Skip to main content

Full text of "Dars e Nizami Darja Sabeaa Maoqoof Alai 7th year"

See other formats


پر ارہ 


أن ایا 


ره وسر ادو 


a 


۹ 


۱ 


7ئ 


نے وو 7 ۰ سر و دہ ہے 
الان اکان ززا ہٹس ھا ام راپ ان غبان 


أنتَرقٰ۔ ح ناري 
2 
OE‏ 


کی لم وار 


ککت اانه 


+ 
اقرا سنا غڑی رط ارھ ی پازار لا قور 


۶ | 
آ ال مجم 
E‏ وز ای ر یر نماد 


3 


ایک مسلمان چان بوچ ےک رق رآن یرہ احادیٹ سول لق اور وکر وب یکنایوں ت یکر نک شو ربھی 
نی ںکرسکتا ھول کر ہو نے والی غاطبو ں کے واصلاحع کے یکی مار سے اوارہ میں تل شع ہام ہے اور 
کک لتا بک طباعت ددرا اغلا کی پرسب سے یادہ اڑج اوررق ر یڑ یکی ہا ہے۔تا مم 
چونکہ بیس ب کا م انا لول کے پاتھوں ہوتا ہےاس نے کرک ی کے رہ جان ےکا امکان ہے۔ لزا قا رہن 
کرام گال ےک اگمراڑی یکوئ ینعی نظ رہ ے تو اوار ءک یملع فر با د ہی اک ہآ نرہ ایی ٹیس ا سکی 
املا ہو کے۔ کی کےا کا م می سآ پکاتضاون صرت جار یہوگا-(ادارہ) 


و اکنا ںکھودنے سے پیلک ای نک ہو چان ےکاعم 
کارب :کا 7مم ۱ 

درخ تک 7م 

در یاوں کے مت روک راستو ںکااحاء 

نرک او رن رکا 7م 

ورو پال لی دوسری نز 7 

صا یں کی وسک جراب 

تہ ر کے بندراور یڑ کک کلت 

السا 


پل کاب نالات ۴ا 


ماپ شر یتو نکیا آ بادکارئی کےا کا م 


احا ےم وات میں لا لن اما مکاکردار 
ا صو موا رمو 

اؤ یک اک با 

زین الا کر وانے کے بعد اوک ےکی مہات 
خی ری چن دتا وصور 

”ایا“ ال سےخایت ہو جا ےگا 

'آ پاد گج ی بکیاز می نکااحاء 


فصول فی مسائل الشُرب 
فصل فی المیاہ 

بم 

الک اقسام 

پا دیرم 

رم 

ام 

ملوکہز ۲ن کےکنو یں اورضپرد ٹیر سے شر ب کان 

ٰ پاے: ور باز وپ فی کان 

لفحم ہو نے کےائد یی کے بی ظریینے ےکا 

تی دوسرے کے پان سےکھیٹر ےھ رکے نے جانا 
فضل فی کری الأنهار 

تنہرو ںکی اقام 

ہر کس سے کید وای ہا یں 


لس یکی ھک میں دوس نوا ںکھوونا 
اد درس ےکنوی کو پاٹ ےکی ڈمدداری 
اذکورہ الا کنووں می ںی کے کم چان ےکا متلہ 


فضل فی الدعوى والاختلاف 
۰ والتصرف فيه 
زین کے تر ربکا وی 
ایز ین سے دوسر ےکی نم رلور وکا 
اخ رک بک نمل 
اخ رک کاکنارانوڑنا 
| ییآ د یکا شمت رک رب ٹل بنانا 


ا انش کشا و وکرم 

اا 

انہرسےاپنے داس ےک ہٹانا 

اش رک نے نب رمتحلقہ زع نیرا بسک رنا 
ارس ریک کے پا ی کارا ست بن کر 

عق شرب میں راخ فت وی رک اظام 

الس مقر وش سے تر ک ادا یی کے لیے شر بک 


اھاب الو ا رور مک اناف 

صرضفٹ ر1 ھی رمت نکی رمل 

ف ان نالف ت کے استد لا لک جاب 

شرا ب کب ہی گی ؟ ابام صاحب اورص انی نکااختلاف 
امام ساح بی دحل 

سک و رت 

مم دروم رش وروی تمل 7 

ربا ست فاط ہے 

کیاشراب ال وم ہے؟ 

شراب ےم ل شدہ ٹیو ں گم 

شرا بو یکی عدادرشری مزا 

بمو رابک 2 

شرا بے تپ رب لکنا 

باذقی ورمن فم 

ایام اوز اگ اوریشرم ری کا اخلاف 

تیر ی شراب لت مرکم اوراختااف 

چو کی شراب ق ال یب اورا کم 

ر کے ملاو دی رین شرابو ں کی تی وخی رھام اوراختلاف 
پا شرا بول کےعلاد ویر شرا الو ں‌کا ا 

امام ابو لوست تل کا ایک تول اورا سے رج 
ا 

وراو راش کے تل ورو شرو ب کم 

لف نیز و ں کم اورعلت 

ندم ویر ھک شراب کےنشہ بعد گ گی اس ؟ 
بے ہو اور کے شالت (۱/۳)شیر ےکم 
پور و شروب مس اختلاف اورولال 


ام شا تی ولٹ ھی کی مح رل عد یٹ ںکاجواب 


سے 


مت 
| پیوس برتتوں مین بنا ےکاعم 
دہ الا رتو ںکی ہار تک ر پت 
شرا بکوس رکے میں تبدی لک نے اعم اورا شاف 
کہ ٢ن‏ جانے کے بعد رتو ں کی ہار تکامتلہ 
اشرابکی درواو رم ٹم 
شرا بک یٹ پینے مدد غر هکم 
اشرا باطو رمل رج استجا لکرنا 
فضل فی طبخ العصیر 
| خصو مق رارک پک جانے کے بعد شی رکا علال ہونا 
ای رے مس پان ما نے کے بعد پان م 
ا نال ے وشاحت 
ام کیئال ے وضاحت 
پیا ہوا پھیشی رر جا نو باق گم 


1 کاٹ الي "ا 


او e‏ بی 


ہاب اجا م شکار کے بیان شیل ے 


|2 تکار جانو ری الیم کےا ایک اسول ایی تر 
اترک دفو کا تو کا ا 
شا ری جانو رجچھوڑ ے وقت ہم اکن نے 


E‏ کا ےک ے؟ 
پل ےو ےک اور 

حرا ت صا ی نکا موتف اورو لای 

بوڈ سارک ما ودک گم 

کتااگرصرفخون بی ےوک گم ے؟. 
شکاراکردہیے کے بح عا ےو ا یکا م 

خا رام ہو نے کی ایک عصورت 

کتاشکارلا نے کے بعد اتی باہو اھا ےو اکم 
زم وشا رل جا ٤‏ فو اس ے کنا ضروریی ے 

اگ جاور س صرف نم بو پائو ری رق باتی موتو اس 
کم 

رت فا یا ےکا 

اگ راتماوقت م کڈ ن کر کاو زج ضروری ہوگا 
فکارک جانو ر کے پر فک پا یں ی اعم 

ایک ہم ال سےمتحددشیا رعلا ل ہو ےکم 

شاپ نے میں خی رکاعم 

وئ سے !نیرو وشک رو ںکا 7 

و نت کیصور تکا تم 

“مو وئ تا نے 

ا موم ما یک کے پ لتو شکاری پا نو رکا شکارکھانا 

گلاکھو سے سے مرنے وا نے تکار گم 

کا ری کت کے اتد دوس کا ل ہا ےکا رکا مم 
دوس اکر زی ہک ےن شکارعلا ل رکرو سے 

77 ات تن کت ای درس سی ری و 


ا 


ر نہیں 
گی روا کی صر ف سادا نکی ہنگار کے با عحث ہوتذ اس 


ارخ٘لفآ ریک یی و خا رسک ہوگا؟ 
فص فی الرمی 
ارخا ےکا سے تی ماراہونو شکارعلال سے 
تارا رواک شاو جیہ 

اک رہ ٹ نی رہشکارکی ہوا پک رھ ل یں ہوگا 
مکی اور پاات جانور 

امک برف کے شکارہونے یا ہو ےک فصیل 
اراس ہف یل با کی موو اکم 


اکر راتظروں ےا وگل ہو ہا ےا اکم 

ایک اشکال اورا یکا جراب 

اجب شکار یل موت کے دوسرے سبب کا اال مونو 
علا لا ہوگا 

ار کے ت کے کے بعد پائی وغی ری کر ےک گم 

خا کے رازن ی چان ےکم 

کد باتع 

بک ےکی ورت میں مر پرتصیل 


برو اویل و یرہ سے شا رگم 
ادھاردار پھر ےفکار م 


اک ونر سے فا م 

ان سا ل می کلام ضاطل 

چم ری ا وار یی کک رشکا رک رنا 

کیا شفکار ےم کل بہنا رور ے؟ 
گار ےک فک کد و ہونے وا فک م 
یی رمل 

برورہ سای پروضا اویل 
اموا اچراب 

ا زیکر یکی پر ردن دع کاٹ دی 
دوشکاری کے بع ردیر سے شکارزی کر 
ایک وضاحف 

ایام ابو لوست او راما مگ رکا اختلاف 

د ور ےشکا ری طا نآ ےک ورت 
مان وا ستل مر ینیل 

| 24 جا اوج 


a 


ران اورکر وی کے اکا سای 


| کن کے کی اورش ری یت 
| ران کے نعقدہونے کل 
| مرون ہے شے پر کی ورت 
| عو تب وط 


شای ر کا جاب | ران کے اخراجچا تی رہوں گے؟ Pm‏ 
رای کاتضوراورا کا کی ارہ ایا ےا٢‏ 
رن پر ضا ےد پ ری کو ہے را نکی تاشت کٹ چ اوراماماویس فکااخلاف | ۱۲۸ 
مرکورہ پالانظر سے اب اشگال اورا یکا جراب اگ رہن اوردی نکی ھت می ل ناوت ہ9 بط لم)یاہرگا؟ ۲۹ 
امام شای ول کی دی ل ای جواب ران کےعلارع موا ےج دخیمرہ کے اخراجات ۲۲ 

ا ردنا پک ای ےک طرف سے نیرداجب اشامات | ۱۲٢۲‏ 
| باب ما یجوزارتهانه والارتهان به وما 
ٰ لا یجوز rrr‏ 
۱ ما کا رک اورامام انی وی کا اختلاف rrr‏ | 
) مشار کے ہکم اوروجہ ۲۵ 
ریک کے پاس رمک ن رکھوانا wl‏ 
ٰ یاس ی شیو کا 4 ۲۲٢‏ 
| زرد مس ےکی وضاحت اوروج 2 
۱ 4 چ ڑکج وی طور سے رن رکنا ۲۸ 


I Phe 


1 


اکر رن پلاک ہو جا نے دی کا تمت کے ائھ کے 
مواز کیا ہا ےگ ؟ 

ایام زفر لپن کا کک اورا نکی ول 

ماورہ اکل تفر 

دن کے مطا لیے کے بعد پل رہن بی کی جا ۓگی 
ملا لی کی ورت یس رک نکہاں می کیا جات ےگا ؟ 

رم نکی فی 

رن نکی ف ری اورد من کی وصولیا لی 

رن دوسرکی چ لو رامات جا ےکی صورت 

مراورہ ل رر 

اک ران کر ہو جا ےوک یاکیا ہا ے؟ 

ران اروخ تی لکیاجاے کم 

رڈ نکی وای کے لیے پپوراد بین وا کر نا ضروری ے 
عقد ہنسح ہونے کیاصورت یں اگ سے 


می ران ۱ یم 
ا اض رہن نی او راک لآ نے نوا سام ۱ ا۲۳ 
| را اکر شخول ہو درستتال rrr‏ 
اتات اورددائَح کے۶ رن درس rrr‏ 
۰ ممونلعیید اشیاء کے بد نے رن درست ے ۲۳۷۴ 
۱ رن پالدر گکاعدم جواز 7 


رن سے فادہا ٹھانادرستگیں ۱ مال مود کےکونش رن جا کی ۲۳۵ 
رخ نکی تناق تکات یک سکوعاصل ہے ا ادرف مش را نکاگم ۳٣۷‏ 
م بی ےر بلاک ہوگیا | کے کش ر در سس Fz‏ 


ا ری اور چا در کے ر۲ نکااستعال 
دوک جا تن کار ی لکا ترک ے 
اکردواھوٹیوں 11 یات ہو 


۱ 
| صرف وم کے رن کے ہلاک ہونکامیان ۳۸ 
مر بروضاحت ۸ 


ْ ےون کی ورت میں ٠‏ ۲۹ 


دوس رک صصور تکابیان اورامام صاح بکی رائے 
ووم ری وج کے تخل رہام ویوس یی کاتول 
صا حب ماپ یکا تا مواط ریت 

رالاق _ 

رآ وروی مر ینیل 

امام زرو کا اشتلاف اوردشمل ۱ 

رم نکی ایک صورت مس امام فر ولویوت تا کا 
وا 


ای رکا رن خودوٹی رک نے 
ایی کے لیے ایارک ن خود رک رتشن 

ایم کے ےرس کے ید نے راان رکا 

امم نیرک ر٠‏ کی ےبچھو نگا؟ 

اکر ا پ ہن رابا ل اپتاقر سے کے بد سے را ر کے | 
اپ اوریسنیردوفوں کے شت رک ترش ےک رین 
اکرو یکارکھا ہوارشن ہلاگ ہے ٠‏ 

ا یروضاحت 

ارت فوزرت بش وی نے اگ رم ارفص بکیا ہو اس 
پم ۱ 
فی ستل وضاحت 

اغب کے بع رارک یکی رور ات میں ہی استعا لکیا 
درام ود تات رکا رن درست ے ` ۱ 

اک کور چز ly‏ اک ہو جا می اوا نکا ۶ 

کشت ر ضا سیت ترمو نے دالا ایک لہ 

ااختلاف میں فرلقن کے دال 

اراک من غل باذع ؟ 

رن ٹیل رکھا لوٹ ٹوٹ چا ےتا یکم 

ا امھ وی کی دی ل کاجراب 


ےت اف 
اور گر 0 رک ےکی صورت 
من می ری چو ںکی ماود وحیشی ت کی نکر 
ایگ ر دو و ں کے 1 
ایے رن کے با اک ہو کا متلہ 
دوش سے اک ےر گن اداگردتۓے کیصورت 
7 او ریک مرن 
و ےتا رن کے دواد د سے 
ان وو لک قارو ےکا سوال 
۱ ای ےت رئن کے ہلاگ ہدن ےکا مت 
۱ فا مکی مو تکی مورت 22) دھےآ و اص ہورگ 
اسان اویل شی نکی دمل 
باب الرهن الذى يوضع على يدالعدل 
اک کی تیر ےھ کے ا رکھنا اورامام ما کک وای کا 
0930 
عادول سے رک نکو لی کا م7 
اکر در رشن پلاک و جا ے ۱ 
را نکا حا ن کس کے پاس رےگا؟ 


ا دوراان یک 
ار نی فرش ی اویل بنا 
امطلق رکا لمت کر 

ارا ئک نکی مو تکاوکالت پراڑ 
درا کی عر م مو جودگی یں رہ نکافر وش تکرنا 

وی لک مو تکا وکالت راش ' 

رپ نکی فی م 

ار کاو تآ جاے اوررا من وج وون مو ھک یاکیاجائۓ؟ 
اوکا لت روط نہ ہو ےکی صورت 
0 

رپ نر شگی کے بعدسی اورکا کل نکی ور ٠‏ 
انس ےکک مان ےب ناف ہو جات گی 

عاد ل ان کے بع کی سے رجور خکرے؟ 

من رمو شت ری کے پا ی موم ٠‏ 

شی نکی وص ولا لی کے لے عادول کے پا دداختیار 

عاد ل کی بیاۓ مرن کے وسو لکر ےکی ورت 
ابی ےش روطت ہو ےکی صورتکاگم 

ام رون فلام کے مرنے کے بح راتان ا ہت ہوا 

اکور وکل برای اشکال اور ا جاب 

| باب التصرف فى الرهن والجناية 


ا 
را٤‏ کے؟ سودوحال ہونے کی صورت 

ران کے رست ہو نے کی صورت ٠‏ 
مشت رک فلا مکی جو یآ زادبی یں امام صاح بکانتطانظر 
فلام کے رن ہو ن کا ار اراورامام زفر وڈ کا کک 
ھرہون لا موہ باورا ولہ بنا 
مرکوروصورت ٹیل راہ نکی تن در یکا ستل 


| ریو ای ہلا کرد ےتا یکم 
دن مو ".01.0 اک کرد ے 


| 
E‏ ر یکو ران عار بہت با 07 
وغ تا 

مر نکا 0090 

عار یت پر کی مون چ کور رکوار ینا 

ْ تی نکردو تمت سے یاد پر رکھوان ےکم 

ار یت پردپے والا دگرتعر مرو شا یکا پابنرکرسکماے 
ا 7720 ۱ 

ست رک مھا ے براورا ست جر ا 
مارت کپٹراہلاک ہو ےکم 

۱ ماخلا فک صورت 

| خرس کےاجراء سے پپیلے ر٢‏ نکی ہل اک تکا ستل 
۱ | عاد یت پد سے دا ےکا ملا موا زاوگرنا 


۲٢۵ 


| 


4 


آم نکی اجا زت کک خر رہ نکوفر وخ کرنا 
می نکی اجازت سےفر وی کے تاج 
می نکی طرف ےک کو ں کر گم 

۱ رم نکی دوسرکی ئن کا کی ر۲ نکی اجازت موتو ف مون 
اووولضوروں 022" 


٢۰۸ 


۳۴۵٤1 


fe 


Pl 


۳۳۲ 


ار نکی رف سے م رہن پر جنای تک 1 
ودنن جات کشا 


کور ہنی لمعقرات صان اورامام صاحب کے ورال 
ات یادہ د ےک ورت یں امام سا حب وشو کی 


|ووروا س 

ادن پر کے فلا مکی تھ تگر چا ےکی ورت مم 
ا ےکور و سورت بی رک کال ہو پا ےکا ستل 
رانک تمت سے دی نکی وضو 

ام رہون فلا کا کی غلام بوڈ ان کات لم 

امام ویو کی یل 

حعخرات rk‏ کول 

اعدم مو نس کون اض لکردرےل دی ت٤ا‏ کیاہوگا؟ 
ام د یت سےا دک ےو رام نک اکر ےگا؟ 

ام دنہ ہاندیی کے ےکم ہنکس ہے 

ایدم رمو ن اپنے براب بال ہلا کر دے تو ا سکم 


ا فصل أى هذا فصل فى بيان المسائل 
| المتفرقة 
| مون ےکانتبدیل ہو جانا 

rr‏ | مر مون چا نو رکا م جانا 


۰ || مہ ونش اضا قاو راف راش ہوا 


م وت لاک ہو جاے اوراف زاش اق ہو ؟ 
م رہوش چا لورکا وو ریم اسع ل کر 
پزگورہپالاسورت می انور موت 
1 مردپ ارد ین ٹل اضا ن کی یٹ 
رکوہ پا سک میں ا کے وال 
| کور و پالا متلہییش ات کے داانل 
I || ۵2‏ 
| رون تدب لکا 
۹ | ستل بالا ہیر شک شرط 


و لے © ا 


گا ہے ج ت 


7 کاٹ نارات ص5 


ت ناب یر زینو لک یآ پادکار ی کے احکام 
| کے یا کل سے 


0 
اح ا ےنت رت TT‏ اض ھسی 
کر یں کن ات نے اکٹ شار نکی بی راگ لکی ےط ر کاب اکر ہے 
بی روہ کے احکام وسات ی بیان کے کے ہیں اک ط رح ا تاب می کی بہت سے سال کرو پک بیا کی گیا مان چ رخو وی 
صاحب بٹایے ا لک تد یکرت ہو فرماتے ہیں وھذالیس بش یک ین جیہ نا قائل نوج ے »کوک ہ رکنتاب میں روہ اود ٹیم ۱ 
کرو ہ کے اکم وسا یک باك ددر د تتا ے ای سے رد جیہ ے س ےک ای میس موا تکا بیان سے اور موات نا ای انا ء ہو ے 
یں او رکا رایت ا نے امرف از رر ان ہے اور اہر ےک زاورا ت ملا سو بان یکی ناقائل 
ھا ہدتے جیں ا لم ان کےا سے سے سا لکراہیت اور کی امیا وات می مت سبت ہے دواو کک ۱ 

دز ۓ پیا روا ایا ہے بای ا۱٣۳‏ وکا انا 

احیاء باب افوا لکا مد ہے ٹس کے ہیں زندہکرنا ٤حیات‏ غا < پال اس سے مراد ز ین وی روک رکاش تکارکی اور 
ق کے قائل بنانا ے۔ 

موات م کے کے سا :اس افو ی ن ہیں مالا روح فیهء ن وہ چ یں میس روح اور چان نو یہال اس کے 
ری ق ہے ہیں پال کی قلس کشر کی وجرے جو ز کل زراعت کے تقائل ت ہو اور د یکو ا ںکا ما یک ہوا ے موا کہا جات 
چ ۱ 

احیاء+وا ت ایک خابت شد ا ر ہے چنا چ د یت پاک میں ے ”من أحییٰ أرضاً میتة فھی له“ یی جم ٹس ےک 
مردہز شی نکوزن کیا( اعت کے لاک بای )و ا یکیلو ہے _۔ 


اھ ھی رواپ وب (EL‏ 


٠.7607 


قال الْمَوَاتُ ينتفع به مِن اَرَاضٍي | لالقظاع المَاءِ عنه اولغكبة لمَاءِ عَليه اوم شب ذلك مماايمتع 


س ۔ 


الرراعَةء سمي بذلك لبطلان ليق 
ترچه: فرماتے ہی ںکہموات دہز ین ےکی سے اتفاں نکیا جا سک ہو یا تو ای کے اس سے یع ہو ےکی وجہ سے یا یی 
کے اس نالب ٢و‏ ےکی وجرے یا ال وج سے جو اس کے مشاب مدان ر وں یش سے جوزراعت سے بال ہوںء بطلا اتا 1 
وجے ٹیا کا موات نام رکا گیا کر 
اللاتُ: 
ينتفع فاده ااا ار اضی زس _ جا نقطا ع )ناء تم ہونا۔ إغلبة الماء پ4 پا کا زیادہ ہو چانا- 

اش موا ت کت ر یف : 

ال عبارت یں موا کی تقیق تک ہیا نکیا گیا سے کا اکل یہ س کک اکر کی زین سے پالی مع ہو جائۓ اورا یکی 
یئ ویر کو م ت ہو یا یلا بآ جاۓ اورز من میس پان ھی ف ہو یاز لن بی ر ت بھرجاۓ یاد یتخت ہو جات ےکا یکو 
جوتنا اور بھوارکرنا شک ہو چا خرضی کی کی طرح سے وہ زان پیړاوار او رکاش کار ی کے اک نہر ےت اسے موا کہا اا 
ہے اورموا کوموات کی ےکی وج یے ےک جس طرع حیدان میت سے اتقا ا یں ر بت ای رح ارضش میید ےکی اف کن 
کی رجا اور اک ھوانے سے اسے موا کہا جاتا ے۔ 


و او رق ی یں بی ہےر اص ے o‏ و ا س 9 رھ ہر سی ھ اس 
قُمَا گان مِنھَّا عاديا لَامَالِكَ لَه أو گان ن مَمَلوُگا في السّلام يعرف لَه مالل بعینه وهو بَعِيد بِحَیْثٌ اذا 


وَقَتَ انْسَان من فی الَْامر فَصَاح اع الضَرّت ذ ب فی 4 فهو مات . 
تنجد: فرماتے ہی ں کہ جوز جن عا وی واو را یکو ہا کک نہ ہو یادہ دارالاسلام می کلوک چو اور ا کا اکر ن ماک معلوم 
ھواورو گی سے انی دور م کہاگ رآ بادگی کےا تر ےکوی انسان جک ییار ےنا ات حا ور مات کت 
اللغات: 
عادى يعدم أقصی 4آ ری )کار ےکا عامر 4آ پاد صاح) چلاۓ ءپارے۔ 

موا ت یکا بیان : 

مورت ستل یہ ےک اگ کو کن ادگ و دیا اوھ ووراکو اک تاور د تاراسم یس کی 
ن ب۲ز کی رت و ی ی ا 5ر 
ا سے ادر چلا کےا ای م۰ کآواز تہ ےا دہز ین موات ےکم میس موک اورا کا احا یکی درست ہوگا- 


1( 2- جلر(م) XETER‏ دج ا لی SILT‏ 


8 0 
1 


mi‏ ژ.- کن ا رھ بے“ ا و و ن3 ا کو ا ۲ Ian‏ ےد رڈ 7ر اھ سام 
قال رضي الله عنه هكذا ذكَرَه القدؤريء» وَمَعنى العادي مَاقم خرابفء والمروي عن محمد ية آنه 


کہہے 2 ٤و‏ را دے رواو 5 ۳ ا روح نی ٹڈ و سے ہ۔ رو وس وار ر ٥‏ ۶ 
يشرط ان لایکونَ ملو کا لِمُسلم أو ذمی مع انقطاع الإرتفاق بها لتکونَ ميته مطلقاء ام التی هي 
رولو 7 کو یي اوو رر ہے وور رد ا 9 و کو رھ و 
گة لملم أو مي تكن مَواتاء ودا لم عرف مالك يكوْنْلْجَمَاعَة المسلمیَْء وهر له مالك 
کے ے سے ہےر نے 9 .0 اس ےر کور ےر مر سح وگریگ کے IS‏ اه پچ 3 ش6 
ترد عليه يضمن الزْرَاغ نقضاتھاء والبعد عَنِ القَرَيَة على ما قال شرطہ ابویوسف تئیہ لان الظاهر ان 
و 7 م ور سے ۶ و و ورو ٹدوڑو بو رور اوہ و ٦‏ ۶ 
ايكون قریبا من القَرَيَة لايتقطع ارتِقاق اَهْلِها عَنه قيار الحکم عليه ومحمد اي إعبر انقطاع 
ازماق آهل القَريَة نها حَقِیْقَة و ِن گان قرا من القريةء گذا دگرَۂ امام المَمْرُوْف بخراهَررا5ة 
سے 3 ۰٢‏ ر ت ۵ئ س سے ا دوو 5 : 
وشم الأئمَة السرخسي اِعَتمَد لى مااختارة ابویرسف تاہید 
زچه: صاحب پداریفرماتے ٹک امام تھ و ری وی نے ایر میا نکیا ے اور ماد کے ہیں جن کا ومیان ہونا فی مم ہو 
اور ابا مہ وشیا ے روک ے کہا مقطا رع ارتفاقی کے ساتھ مات ا کسی مسلران اڈ یکا لوک ہونا حشرط ےت کے وہ مطلقا مردار 
بوجائۓ ء ری دو زین چ ی مسلمان پا و کموک ہو وہ موا تک موی اد راگ اس کے مان ککا پید نہ موز دو اعت امین 
کے لیے بو او راگم را کاکوکی ما کک تاچ مو جا ےلو ا ںکوواٹی کروگ جات ۓےکی او رکاش تکاراس ےنقصا کا ضا ہہوگا۔ ٠‏ 

اورامام قد ورک تل ن ےآ بادٹی سے دور ہو ےکی جو با ت بی ہے ددامام ابو لوست ول کی کا ہوی شرط سے ای لی ےک 
کا کی سک رجز کن ی سے قریب ہوگی اس ز یکن سے ابل کااتفاں نفٹع یس موک لی زا تر ب کی کا بار ہوگاء اور امام 
مھ جیپ نے اس ز مین سے مق ایی کے اتفاںع کا انقطا مجر مانا ہے ہرچن دک دہ ز ن ”فی کے قرب ہو اییے بھی اسے امام 

خاپرزادہ نے ییا نکیا ےکن اس الانم یا نے امام ابو لوست وپ کے اتی رک وقول پاتتا رکا انا رکیا ے۔ 

اتی و 
اللغات: | سے 
طخراب )»ويا [قدم پچ پان ہیا مو ۋارتغاق € اٹھان۔ يدر مدار ہوگا۔ بإقرية 4ت ۔ 
آم یفک عپارت میں قودا تک لوج : 

صاحب پرایرفرماتے ہی ںک موا ت کی جوتھریف اٹل یس بیا نک گی ہے ا کو امام تد وری ولٹھی ےکی میا نکیا ے الہ 
ال ٹس فما کان منھا عادیاکی جوعبارت ہے اس میں عاد یکا ہوم دک بی ےک دو ز ن سکا وران اور جج رہونا ترم ہو چا 
ہو ہکفابی شیل ےکس بن مہا مات ہک ر ہے اسے عاداور اوی کے ات متص کر تے ہیں ہ رال قد ورک یں لو موا کی 
وی شی رک ی ہے جو اس سے پیل دالی عبارت کے تحت بیا نک گی من اما مہ وخی نے اس ٹم اس شر کا بھی اضافہکیا ےک 
دات ووز ےجس سے لوگکو ںکااشفاع تح ہواور وہ ز نعصسی سلبان از یک یکھلوک نہ ہو جاک دو می مطاقے ہو جا ۓ اور 
چوک عد ی ”من أحیی ارضا میت الخ“ س می یراق ا نکیا گیا ے ای لے المطلق إذا أطلق یراد به الفرد الکامل 


ا7 بل جلرزع) EOL FIER‏ ریو ںآ بادکا رکا کے اا 
وانے ضا لے ےچ راس ے می دکا فر وکا ی مرادہوگا اور می کا فر وکا ی بی کو وی ملمان اذ یک موک تہ موہ ای لے 
امام مھ وی نے موا تک یی می اس شر کا اضا کیا ےہ چنا نی اہ وہ ین لدان یا ی مس سے کی کیاوک موی تو اک می . 
کیامفبوم صاد نی لآ ےگا اورا کا احیاء درست کس ہوگا۔ 
وماذا الخ فرماتے ہی ںک اگ کول ومان ز ن اسک ہوکہ اس کے ماک کا پع ی نہ ہو اور نہب یکول ا کا مدگی موز ای 
سورت مل ووز ین اعت این کے لے ہوی اور ری س نے اس زین م کاش ی کار یکی اس کے بح دای زی نکاکوئی 
وارث کا مر موا لو وہ ز یکن اسے دے دکی جائے کی وکا از ے ان ن سے ج یع اٹھایا وگ اس کے ابت در ما کک اٹ کو 
تاوا ند ےگا اک دج الکمال دہز ین ما کک کے پا وای یکروک جائۓے- 
والبعد عن الخ ا لکا اکل ہہ ےکہاس سے بین مس جو وہو بعید عن القریة کا گم میا نکیا گیا ے وہ دراصسل 
امام ابو رسف وای کی شرط سے جواھوں نے موا کی او ی شع کے سات کا ے اور اس شر زک عل مہ با نکی س ےک ہموات 
کی اصل عل انقطا ‏ ار تھا وا تار ے او رآ ا رک سے دود ہو نے ا ریب ہونے پر بی اظفاع کے انقطائ اور عم انقطا کا فیصلہ 
ہوگا وک اہ رآت می بک می آر ا ےک جوز مینست او رآ بادہی سے قر جب موی اس سے امل یکا اتفاع ع یں ہوک الد جو 
ین ات ورک ای ے اظفاع ع ہو جا ےگا اک لیے ہم نے (امام ابو پوسف ‏ قرب اور بح دکوعلت موا تقر ار 
دبا ہے اراک پیم ]شی زین کے موات ہونے یا نہ ہو ن کا دا ہوگاء اس کے برخلاف اما مک وی نے ا اع کے انقطا رح اورعدرم 
انتطائ رک دارراے چنا نگ رکوئی زین “ی کوزن E‏ سے الیک اتی ع تلق مولو دور ہو کے پاوتودوہ 
زین موا نیس ہوگی ای طررح اگ رکوئی ز ن ی ےقریب ہکن اس ے ال ایت یکا اقا شع مونو قریب ہونے کے باوجود 
دہز مین موا تلبلا ےکی ال سے معلوم ہو اکاک علمت اشقا اورعدم اھا ے اور بی امام بن این خوا ہرز اد ہک کی راۓے 
ہے او دی ای و کک امام ابو لوست انی کی بیا نکردوعلت او رش راو شس الام ری بھی ایا رکیاے۔ 


O. 2> و دروم کیک 2 ا سو ری‎ f وی ںہ‎ ELE 
ٹم من احیاه بان الامام ملکةہ ون احیاه بغیر إذنه لم يَملكه عند ابی حَيفة معي رَقالا ملك لموله اقا‎ 


س ۹ج ۲ و سا ھا و وہ کی ر 3 7 ص سرا ص ظا رڈ“ 2 جع ے8 

ص0 وله یه 9 ((لیس لِلمَرْءِ إلا مَاطابَتُ به تفس إِمَامه)) وَمَا رََيَاه يَحتَمل انه اون قوم 
أ م گور ریہ م #7 دے در , اد سی ہہوے م ٤ور‏ 
لاتصبَ شرع» ولاه مغنوم إوصوله إلى يد المسلمينَ بإيجاف الخيل والر کاپ فليس لاجر ان بحص 
به دون إڈُن الامّام كما فی سَائِر الْعنَائم. 
ہے ی اط اک کي کا ااا ا 
ڑچ : پھر تس نے اما مکی اجازت سے موا تکوقائگل اتفاع ہنابادہ ا کا با کک ہو چا ےگا کین اگ رادا مکی اجازت کے 
فی نے موا کو زنر وکیا ق امام ابویفہ ایا کے یہاں دہ ا کاک نیس ہوگا حرا ت صا ین الا فر ہے ہی کید مالک 
ہو جا تۓگاء اس ل ےک ہآ پیک ارشاد ےجس نکی عردوز می ننکوآپادکیا تو وہ ا یکا ہے اورا لے یک وہ ال مہاں سے 


رد کے ود کے سے Of“‏ ے 9 وع ا برد ار .. د 0 ےگ فو 
((من اخیٰی ارضا ميتة هي )) ونه مال ماح سَبقَّث يده اليه قيمْلكَةُ كما في الطب وَالصَیْدِہ ولابى 


أ AGRE S8‏ رن ک7ا ےا 
بن یکی طرف اس کے پا تھ نے تہ لکی ہے لپا دہ ا کا ا کک ہوگا ی ےکی اور شنکار ٹس ہے حضرت امام اب وینہ ٹہ کی نل 
آ نأ کا ار شادمتقدیس ہے انسمان کے لے وجی سے ہے اس کے ادا مکی پئ کے اور وہ عد بیث کے حرا ت صا ین بنا 
نے یا نگیا ہےاس می اال س ےک و ہک ناآ م کے لیے اجازت ہو اورشر ا لج تک قر رنہ ہو اوراس ےک یک مال نیعت 
س کون یگھوڑوں اوراوننڈ سکودوڈانے کے تھ می بیز مین مسلمائوں کے پت مکی ہے با اما مکی اچازت سے ارک یک یگنن سے 
لیے اس کے اتی شل ہو ےکا دل ہے جی ےک اغنام میں ی یم ے۔ 
اللغاٹ: 

طاحیاہیہ ا کو زند ہکیاء قال اھا نایا۔ لاِڈن پچ اجازت۔ طاسبقت ) بل ٹیا ہے۔ فلا حطب )چ ایی نکی 
کگڑی_ إصید 4 شکار۔ طاطابت بی خوش دل سے ہو۔ طایجاف 4 مشفلت د ینا تا إخیل کو ڑا 
O‏ رواه الھیٹمی فی مجمع الزوائد ۷/٤‏ و البخارى فی الحرث والمزارعۃ والنسائی في السنن الکبریء 
رقم الحدیث: ۷. 
9 رواہ الطبرانی فی المعجم الکبیر ۲۰/٤‏ برقم ۳۵۳۳ و في الاأوسط ۲۳/۷ برقم ١۷۳۹‏ عن معاذ نش . 


احیاۓموات س اذ ١ا‏ کاکروار: 
TR‏ نے اا مکی اچازت اوراس ےم ےکی وړا اورت رز نکوزراعت وغیرہ کے اٹل 


نایا تب تو پالتاق ووس ا ںکاا تک ہو جا ےگا مین اکر اما مکی اچازت ےا یش نے ار ھی ےکا احیا ءکیا ایام م وٹ 
کے بال وہ اکا مال ک ہیں ہوگا کان حعثرات صان ےجا کے بیہاں اس صورت یل کی کی اکا ما تک ہوجاث گء ان 
را تک مل ہہ ہ ےک ہآ پان ایک موق پرفرمایا من أحیی أرضا میدة فھي لہ کس تی نے سی مردہادرتجمرز ۲ نکو 
تاک انقارع تایا دہ ال لک یمملوک ہےء اس عد یہ سے ان حرا ت کی دوجراستنداال اس طور ہے س کرای حد یٹ یل مطلق احیاء 
کر سے وا ل ےکوز شی کا ما کک ہنایاگمیا ہے اوراما مکی اجازت اورا ک ےم مک یکوکی راح کیل ہے اس ل ےک ابا مکی اجازت کے 
اش بھی ایض نے موا کا احا کیا و کی وہ ال کا ا تک ہو جا ےگا 

ان فرا تک شی وکل ےس ےک اش می ایک مال مباجع ہے اور مالس مباج کے تاق ضار ےک ج پیل ا قبضہ 
کرنے وہ ا یکاعملوک ہوچاتا ہے جیے اگ رکو ی س جنگل می ںآ ی اور شکار پر جن کر نےتذ اما مکی اجازت کے بی بھی دو اک 
ماک ہو جا تا ہے اک ط رح مورت مت یں کی اما مکی اجات کے بی ھی ار می رکا احیا وک نے دالا ا کا ما کک و جات ےگا- 

ولاہی حنيفة حضرت امام ا م وای کی وکل ے عد یٹ ہے لیس للمرء إلا ماطابت به نفسھ ن انان کے لیے 
وی ال لین کان ہے ےسے ا کا امام سے پین رک کے دے دےء اس صحدیتث سے وجہاستقل رال اس طرع سے ےک اس میس 
اتات ال کے لیے اما مکی پئ ہاور اس کے انتا کولا زی قراددیاگیا ہے اود اتا رازن سے ا کے در ےکی جزز ے پاک اام 


ai‏ سو وو پا عو 
ایا 0 کا احا کرجا ےا وو ا یکا ما لن کی ہوا 

اس لی ےک لعف وکل ہہ ےک موا تکا احیاء الست ہے یوک یز جن پیل مت کن کے قیضے می تھی ران سے 
ملمانوں نے ج کک ر کے اورکھوڑو ںکودوڑ اکر ماک لکرلیا ارامہ مال أیمت ب کی اور ال خأنیمت کے تلق ضا ہے ےک اما مکی 
یں ر یاوس ا کا ما ایک ٹیس وکنا ای ط رح صورت ستل می بھی ادا مکی اجا زت اوراس ےم 
کے بخ کو شی موا تکا ما کک یں ہھکتا۔ 

ومارویاہ الخ فرماتۓے پک حطرات صا یں ہیکت ے جس مد یت سے اتر لا ل کیا سے اس می کی اخال ہیں اورینس 

رم ال عدریٹ ے مطات کک کا ہوم تک ر ہا سے کی طر ہوم کی تکل ر ا س ےک میا جات عام ت ہہ بک کی نیا قوم کے 
لیے ہواورش بجعت ںی چگ اس طرح کم وارد ہے چنا ایک مو بآ پا نے فر ہا من قعل قتیاڈ فلہ سلبہ“ نی جس 
ن ےک یکاف کو ماردیاا ںکا اباك ۷ار نے دا ےکا ہے میم عا میس ہےہ بک ای یکو قو م کے لیے ے اک طرح ورت مک م 
ھی من أحیا أرضا متیة فھی لہ کمک یصو ی قوم کے لے ہو ےکا اتال ے اور جب بعد یل ےت رای سے 
استرلا ل کی سکیا جا عا »کیو ضابطہ سے اذا جاء الاحتمال بطل الاستدلالء اک طرح حضرات صا یں بیدا کا سورت 
ستاو طب او ریش پر قا سکرنابھی درست کی کو رطب اوش می لب یھی اجازت اما مکی ضردر یں پڑ لی اورنہ 
ہی ان شی امام کے لی کسی تا نشی سکو ما اتک :نان کان ہے می وجہ ےکا امام ن ےس یکو طب او یش نکی اجازت 
ری اورا سقس کے جح کرنے سے پ کی دوسرے نے اس مر یرلا او وزطب رض صرحاھ ی 
ان رولوں رورت ست للوق ںکرنا و ہے۔ 


ا 7 و پت 3 سر . ت ص 3 ي 3 7 کے و یت ہج 2 ت تپ e‏ 

َیَجب فيه العضر لان ايتذَاءَ تو ظيف الخرَاج عَلّى المْسلم لیجوزْالا إدا سَفَاه بمآء اناج لان جيل 

دو و وپ2 س٦7‏ 3ئ 7 ہو ر کہ و نر دو رٹ و دو ہے پل پیر لے ت ت 
يكون إبقاءَ الخرّاج عَلى اعتار المَاءِء فلو احيَاهًا ثم ترکھا وَرَرَعَھَا غيرة ققد قيل الثاني أحَق بهاء لان 


ا ہے کو کم کے کک ھ ور کے سے ح۔ جا ری 0 ہج رک وی کت رہ 24 ص و 
الال مَلَكٗ إستغلالة لارقبتها قاذ تر کھا كان الغانی اَحَق بهاء والاصح ان الأول يترعها من الثاني لانه 


رطف اب ر2 را ی ا ا ر کے ےو 9 دو ر 2 رو رگ و رر 

لها بالاحَیاءٍ على مَانطقّ به الحَديث» إذالإضاقة فيه بلام اميك وملك لايرول بالترك وَمَنْ أحبى 

کو گ2 رو ری 7 2 5ر د ا 9 9ے سے 2 7 ر نی لڈے 3 3 

ارضا ميتة ثي حاط الاحیاء یجوانھا الاربعة من اربعة تفر على التعاقب عن محمد رون ان طریق 
:7 ۲+ 27 2 

ر 1 ت2 و 9 2 یب جج 0 0 مر چ ھا 

الاول في الارض الرابعة لتعينها لتطرقه وَفَصدالر ابع إبطال حَقه. 

سکیا : ادر اں شر داجب ہوگا اس ےک لدان پرابا وخراع قر دکرنا ہا یں ہےء الا ےک جب اے خر اتی بای سے 

تاداس سل ہک ای وف ت خ ار کو بائی دکھنا ای کے اختبار بر ہوگاء بی راگرز می کا ایا ءکر نے کے بح داسے چھوڑ دیااوردوسرے نے 

ان یش می کہا گیا کہ دوس راشصص ا کا زیادومقترار ے اس لی کہ پہلاشھص اس ز می نکی پیدادا رکا ما تک سے ہکا یکی 


9 021 جلر(م) LATE DSTO‏ زسااملعو ور 
زا کا لپا جب اس نے مھوڑ وی تو دوس تنس ا کا تی دار موک کان ا بی ےکہ و ےکلہ 
احیاءکی وج سے دہ ا لک ا کک ہو چا ے جیا کہ عد بیث پاک نے اسے میا نکیا ہے ال ہکا می لا م لیک کے ات اضاقت 
ہےادرسچھوڑ رین ےرگ یک طت زا یکین مون 

ٹس نے سی مردو زی نکاا جیا کیا اراحیاء نے ال کے چا رو ںکوفو ںکو کے بعر یکر ے چارلوگو ںکی طرف ےگ رلیا 
ت امھ ول یڈ سے مردبی س ےک پیل س کا اک ی کک این سک ات کے تن ےعالا ںکہ 
ےکن نے ان سیق نک اف کر نے کا کیا ہے 
الات : 

فڑعشر دموا ل صہ۔ جو ظیف امت ردکرناءلاز مکرنا۔ اسقاہ ‏ ا یوسرا بکیا مو۔ إ(استغلال پ4 پیراوان مل 

آ دن فاتطر ق چ راست بنانا۔ ۱ 
محصول موا کش رہوگا: ا 

ورت مکل مہ ےکہ ج ب گی ادان نے ارت می دکااجیاءکیا ای زم نکی عاصلات ٹس سےمسلمان کشر داجب ہوک 
کم چا سے پیا شی را قرر تا ای س لان رای ین می قرات عق کر چا یں ہے ای لے اس 
کشر تی واجب ہوگاءالہت گر اس ز می نکی جیچائی خر ای بای ےکی کی ہو بچلراس میس ابا ھی شراخ واج بکیا چا ککتا ے × یوک 
ال صورت میں فراع مقر رکرنا پا کے اب سے موک اور ارا یکی موت پا لی صر موی ے ای لے مہا ےکرام نے باش 
کے اف دد یا کے پافی اورسحنعدددظیبرہ کے بای کے اتتبار سے زیمیتو ںکی پیړاوار شش ا نک الیگ مو مت تا مکی سے ای ط رح مورت 
منلہمی گی ارز می نرا ھی پا لی سے کین گیا ہو2 اس ٹیل فراع داجب ہوگا۔ 

فلو أحیاہا الخ ا کا عائگل ہے ےک ریس نے ار می ےک اہ وکر نے کے بعد ا ے یوڑدیا اور اس می کا شت 
کا ویر واش کی نی دوسرے نے اس می کی کرک اب ای زی ن کات کون ہوگا؟ ہلاس ما دوسرا؟ صاح کاب 
فرمات ہی ںکہاس میس دلول ہیں 

(۱) پلاقول جوفتہابواا کی وڈ ای کا ے ہے کہ دوسا نس اس زی ن کا زیادوحترار ہوگا 827 انس اس فی نکی 
عاصلا ت کا ما لک سے کاک کے کین اور ذ ا ت6٤‏ اپا جب ای نے اس زک نک وچھوڑ وی ادر ا لکاش تکار ی یں کی ت ظاہر 
ےکی کاش تکار یک وتی ا کا کک کی ہوگا_ 

(۴) دوس تول جو عابت شا اور اخ کین ےک A DE‏ کک کی موگا اور 
"9" و e‏ ےء یوگ اک نے اکا احا ءکیاے اور صد یٹ ”من أحیی ارضا میتة 
فھی له“ ٭ یلا شتی کے و میگ کی طرف ا کی ضاف یکی سے ای چو یی اکا کک کی چک اورک مرچ جکر 
EAI‏ حا ار ارت تک زی کیو سا E‏ ءا لیے وڈ ن ےکی ہے دوس 


0 الال جلررم) ال ےت نے ےا یا رزمینو ںکیآپادکا کی ےا 
ای زی نکا ما لیک یں ہوگا۔ | 

ومن أحيى الخ فر ات ہی ںک ای یں ےکی زم ن کا احیاکیاال کے بعد کے بعد کے چارلوگیں نے اس ذ ین 
کے پارو ںکوفو کا احیا کر کے ا کا اما طکرایا تو اس سیل ہیں اما کہ ول سے مروگ س کہ 27ہ راستہ چو ج ےکی زین 
یش ہوگا وتک جب پیل مو ںکناروں کے احیاء کے وفت وہ نامو ر ا تو اب چوا کٹارہ ای ےرات کے لے کن ہوکیا 
72 نے ا کو ےکا احیا ءکر کے ال کا راستہ بت دکرن چا پا سے اس لیے ا لک ہے چا ہت سود موی اورا کی کی احیا مرگ ردہ 
زین یں پیک کا راس گا اس نی ےکا لک زین یلین کے رات کے لیے تین ہے۔ 


و 


سے رد نے ا دم سے ےد ا ٹو9د ھ9 کچ خ در ےو 33 ٤ی‏ د ۶د وےے الد 
قال ویملکۂة الذمي بالإحياء کم یملکكة المسلمء لان الاحیاء سَبب الملك ن0 ان عند ابی خیفة ا 


اذ الما من سرطه قیسُتویان فيه كما فی سائ اباب الْملك ختی الإستيااء على اصن . 
زچه: فرماتے ہی کی رح مسلمان موا تکا مالک مو جانا ے ای ط رح د یکی امیا ہک کے ا کا ما کک ہو جات ےگا کوک 
احیاء کی تکا سبب ہے :لین امام ابوعیفہ وی کے یہاں اما مکی اجازت ای کی شرط ہہ اپا لان اور ذئی دونوں کک میں 
مساوئی ہوں کے جییے دنر اسباب ملک شی ہو تے ہیں یہا ںک کک اتیل کی جما ری اکل کے مطا بی (مساوات ے ) 
اللَات: 
ٹیسحویان ب4 دوفول برا ہو تے ڑں۔ فاستیلاء کچ تش 

یکا ا کک جا: ) 

مورت متلہ یہ ک جس ط رع ادن می رکا ایا ءکر کے لدان اک ما کک ہو چات ہے ایر رکو زی کی خراب اور 
دبیان ز ش۲ نکوقائل اتا بنا نے نو ووی ا ںکا ا کک ہو جا ےگا کہوکگے احا لیت بب ے اورسبب لیت میس سک اورزی 
دولوں مہاب میں لپذاجب احا م ےن میں مکی کا مبب ہے تذ زی کے می ںبھی یی کا سبب ہوگاءاورایک زی بھی اجا 
موات سے ا لکاما لک مو چا ےگا الہ تکیت کے لیے امام صاحب رای کے یہاں جن سط رس مسلم ےکن میس اما مکی اجاز ت شرط 
ہے ای رح ذئی کےا بھی بہاجازت شرط ہوگی اور اچاز ست امام کے اب راحیامءکرنے سے ذٹ کی ار می کا مان کیل ہو 
تاراما مکی اا زت سے اجیاءکرتا ہے دہ ما لک ہوجاۓ کا »یوک ای کے جن می بھی سب کک پیا گیا ای لیے ھار اور 
ڈیو ںکی بی سماوات استیلاء مم بھی ے میتی جن ط رع اگ ملا کار کے اموال بے تال بآ ہا یں تذدہ ان کے ما نک ہو جاتے 
ہیں اسی طط رب اکر زی اورکاٹر جعارےاموالل پا ا بآ جا شی تو دان کے مالک ہو ہا یں کیو سبب لک شی اتترا میں سم 


اورک فردونوں برابر ہیں - 
کے د رر رر کو پک رس کک ۔ و ف ا 3 ابو ہے بر ہہ ت س 
فال ومن حجر ارضا ولم یعمرهًا ثلاث سنين اخذها الامام وَدَفکھا إلى غیرہء لان الذفع إلى الاول كانَ 


رد رو و 9 9و 9ے و روو ڈ سس ور رر ”د 


ام و سے ہے 7 - ےت نے 2 رو تے دہوں : بر و 
ليعمرها فتحصل المنفعة للمسلمين من حَيث العشر وَالخراجء فاذا لم یحصل یدفعة إلى غيره تحصيلا 


و ۰ 
اٹ اصع جرم مد مور QILÊ ORI‏ 
لقصو ون ایر لیس ياخُیاو مله یہن الإخْیاء الما هو رة وَالَحْچیر ولام سی 
بردتم او موتا وضع اجار حول اماتا لجر غرم عن ابه لی عر ملول ما 
سے م 9ے دو 8ہ یں کے ہہ @ ۶ء رال تر وو د ln‏ 
گان هو الصجیح» ونما شرط ترك لاثِ سین قول عمر زد لیس لِمتَحَجر بعد َلاثِ سيين حَقء 
م Itir f‏ 3ت 3 3 و سے سر می اس اوور fs,‏ سے مر .7 ا د 9 
رد عْلمَة لاڈ مِنْ رَمَان زجع فيد إلى وَطیه وَرمَان يحَصّی مره فيه ثم رمان زجع الى مَايَحَجَرَة 
رد وی د ظ5 7 با 5 ر وو ر م سص ہو رو و 
دراه ثلاث سيين لان مَادُوْنَھَا من السَاعَاتِ راليام والشهود لايفي بلك وادا لم يَحضر بعد 
و ا E‏ ص رو 7 7 ای 1 1: دوے ےر 7دا و دو 4 1 
انقضائها فالظاهر انه تر گهاء قَالْوٰا هذا كله ديانة ما ادا أَحْيهَا غَْرَ قل مضي ظذہ المد ملکھا لتحقق 
ةدود اول صَارَ الاسام ق بره وأو مَل ہرز اعقدُ. 
تڑچه: زاتے ہرم رٹ نے زین مس بتر کا اورشن سا کک اس ےآ بد سکیا تو ام ال ننس سے زین نےکر 
دوسرےکودے در ےکلہ ف LENE‏ گات سل رانو ںکوفٹ اور تراخ کی فصت ما اص ہو مان جب 
نفعت اسل نہ گی تی ل لقصو و کے لے امام کین اسے دوسرےۓکودے دےءاوراس لی ےکی اح پیل کرای کے 
ذریے ا کک ہواجا ے یرتک احیاءا آ با دکارئ یکا نام ہے او رکید اطلام کے لیے مو ہی اود اعلا مکا گر ای لیے نام رکا میا سے 
کوک ای عحرب موارت کے ار وکر ویر رک نار تے کے یادوصرد کو ای کے احیاء سے درو کے کے لیے ایی اکر ے گے لباووموات 
یلک می رباج اکہ پیل تھا بی ے۔ 

اورامام تہ وری ویر نے تین سال چھوڈ ےکی شر حر ت کے اس فرما نکی وچ ےل ےک پرا نے وانے کے 
لیے تین سال کے بع دلو ن یں ےء اور ای ل ہک جب اس نے اس پرنشان اد ی تد ایک ز مان ےکا ہونا ضرور ی سے جس شی وہ 
اپ ون لوٹ کے اور ایک ایا زمانددرکار ےجس میں وہ امور احا مکی تیار یکر کے پک روہ ز ہا یں بر ایی چ رکردہ ز من 
ٹش وای ںآ کے ہمارے اندازے سے جن سال ہے کیونکمہ اس ےگ جو یں ہیں اور ایام وتچ ہیں دہ ا کم کے کان 
یں ہیں :کان ج ب تین سال باہو نے کے برک ونس مارد ہوا ظا ہ رمیا ےکا نے ا ےمچھوڑ دیا ے۔ ۱ 

حطرات مشار نے فرما ا کہ ہے د اتتا ےکن !مرا ممت ( ہی سال )گے سے پل ےینس نے ا زک 
اتا کرلیا تو وہ ا کا مالک ہوجاتےگاء ای ل کاک طرف سے ایا ہق ہے ن کہ پیل کی طرف سے لپا ے ھا پہ بھا کر ےکی 
طرع ہوگیا ہکیوکہ ہیی کر وہ ہے تا ماگ ررکی ےک را تو عقد ہا ت ہو ہا ےگا ۔ 
اللغاث: 

حجر پچھروں ےنٹان لایا۔ ولم یعمرھا) ا کو پار ںکیا۔ فإ إعلام) اطلاع دینا۔ إیخصی 4غا 

کر سے شی نککرے۔ طالایفی )۲ کن ہوا ے۔ ا نقضاء کر ر جاناشتم ہونا۔ ل استیام )رٹ لاء بھا و دینا۔ 


3 انال بر اھ اب سے EOE‏ یتو ںکیآپادکارکی ےکم 
٭ روہ ابویوسف فی کتاب الخراج باب احياء الموات. 
ز مین الا فکمروانے کے بحآ پا رک ےکی عبلت: 
صو رٹ ستل ہے ےک اک ریخ نے ارس پیر کے ارگردپچھراورآیینٹ ویرہ لگاد ہے او تین سا کی اس می کی اور 
کاش کا ری کی لو تن سا لگنذرنے کے دام امین ای زینک کور سے ےکر دوس ےآو د ے دے »کوت اس 
زع کی ناق ےی )لدی چان ےک وہ ا لکا احیا کر کے اس می ںکحیتی ویر هک ے اود ا یکی پیدادار ےتشر اورش اخ 
ویر ادامکرے اور اک سے دن رمسلمانو کو قا تدم حال ہو ہلان جب اس نے صرف چہار دلواری اکر زسم نک و چھوڑ دی اور ای 
یق ور و ں کی تلا ر سی ےکہاس زین سےمسلمانو ںکوکوئی فا تد ہیں ہواءاس لیے امام ا اک پاب ےک تفع تو مس کی 
سے ےی جج ئا یس سے نہ 
۱ وک یکھاۓ اورمسلما نو ںوھ یش رو خی رد ےک رکا ۓ _ 
ربا ست پیک کات چوک ای نےصرف پر ایا تیا اور ر ا ائمنٹ لگا نااضیاءئیل ےک ای سے کیت خابت ہو یرتک 
احیاملؤ 7ے ٥ز E LSE E E‏ 
موات کے احیا کم ہو ہاے اور دہ ای زین کے احا ء کے تلق و سکیس پرا ای سے اناا نکا ایا ا تقصو دق سل ہوگا ان 
کین اور سلمومقمودعا میں موک ای لے دوزم جی یر سے پیل فیا تی ای طرں گی ر کے بی کی فر ملو 
ر ےکی اوردفسر ےآ کے لیے ا یک احیارکرنا درست اور چا کہ ہوگا۔ 

وانما شر ط الخ اک ماگل ہہ س ےک امام قد وری ویر نے من میس جو ین سال تک چو ڑ ےکی شرط کا ے وہ 
ورال ححقرت فاروقی م کے اس فرمان گرا ھی سے اخوذ ے جس شل آپ نے یہ ارشادفربایا ےک لیس لمتحجر بعد 
ثلاث سنین حق ےکا سس لس ا 
اتا رر ےگا ال رگن ال انان روما کر ا ےآ بادکر لیا ےل یک سے وریہ امام این اس ذم نکودوصرے کے جوا نے 
کرو ےگا 

ولأنہ الخ فرماتے ہی ںک ہن سال کک اننظاہکرن ےک کی وکل یہ ےک ہوسا ہے دارالاسلا مک رقبہ یڈ او اور ا کون 
ا مرا ےکی دوردوسر ےکنارے پر ہو اہر ےک نان لگانے کے بعد ایک ایی 0+ 6و سض 
اپے جن جار وای ںآ کے اوراحیاء وآ بادکار یکی تار یا ںکر کے وکن کہاسے اغ ون جانے میس یک سا لک جاۓ اور 
دن سے پیدرل کلک رآ نے میس ایک سا لک جائۓ اود ایک سال احیاء اود امور احیاء ک عم وا تام یش لک جاۓ ١اس‏ یکل 
تن سا لکی دست درکار موی اور اس ےکم کاز مانہاحیاء کے لیے نا کان ہوگا لپ اگ تین سال کے اندر انہر وو کر اح کر لتا سے 
تب و اس زین پړا یک ت بتر ار ےک یکن اگ رین ال تک ووک ںآ تا ہے امام سلمی نکر یر اختار موک کہ دہ سے چاے 


7 “+0 لر EAGLE SR SOX‏ ئن 
ہج ےت جو رت 
قالوا هذا الخ و رت ھب EE‏ 
کک کے بر تمن سال سے پل ہی کو ی ا ے؟ پک رکے اس می کاشتکار یکر لے وہ ایک ملو ہوا سے 
٦‏ یش 9 ء ایا گیا سے اود عد مث ”من أحيى أرضا میتة فھی له“ کے خر مان سے یکو ارس میرک 
مالک تراردیا گیا اپا جویی ارش می کا اجا نے کنا تک ہوگا اور چون گر سے احا کات ہیں ہونا اس ل مجر 
اا یں ہوگی او ری کے بعداحیا کر اکٹ کے بھاپہودسرے کے عا کک ری ادد ھا ھا ا 
اکر چ کروم ےتا ہم1 اک رکوئ یٹنیس ایا کر کے عق رک لوا ےا عقد ات ادر درست ہے اک ط ررح ورت متلہ می بھی اکر ی 71 7 
کے بعد تین ال سے لے احیا ےکن اکر وہ ےتا م ای اکر نے ےگ اشن لکخریرموجاۓگا۔ - 


a‏ د دودو وو د او ور ہے 


ثم التحجير ديون بير الْحَجْر بان عَرَزَ حَولهَا عصان يابسَة أو فى الأَرْض ََحْرَق ايها مِنَ الشُوْكِ 

أو حَصَة ما فيه مِنَ الْحَفِيْہ ن ارشرہ وله را کر کرت عا غ ا 
لیمتیع الناس من الخول أو حَفَر مِنْ بير ذراغا أو ذراعَينء وفي الاخیر ورد ابو 
زچه: پچ یوی پچھ کے غ ےکی ہو ہے ای طورکہز مین کے اروکرد سوک یککڑیا کاڈ و سے یا می نکوصا فک کے اس ٹیل جو 
کے ہوں لیس جلادے یا قح لوان ا کا کاٹ دے اور یں ز مین ےاروگروڑال د ےکن بت رمل گر ےا کہ 
لگ اس می رال ہونے سے باز ر میں با ایک دوپ ت کنوا ںکھودرےاورآخریی صورت کے تا مر ۓ واردہوئی ےر 
طانحجیر بک روش نان زدہکرنا۔ إغرز4 گاڑ دے۔ طڑاخصانپہ شہنیاں- یابسة4 خنگ۔ 
طانقی صا فد ے۔ طاحرق پچ جلادے و حشیش 4 ج کی بوٹیاں احفر کھوردے۔ 
ےک چن رما صو رت : 

صاصب اہی فما سے ہی ںک رگ کال صرف پٹھ کے ساتھ نا نہیں ہے 2020 E‏ 
نکڑیا ں گاڑ یں یا زی نکوصا فک کے ای می ج وکا ے تے ای جلاد یا یا زم نک یگھاس پچلاکی او رکا کا کر اسے چاروں 
کناروں پر ڈال دی اور کرای کے او یی ڈال دی تک لوگ اس زین می واف نہ ہوں تو یہک گر ےلان داش رہ کہا 
صورت میں کی ڑا لے پر اکتقاءکرے اس کے عطادہ رشن ک ےکزارو کو بہت زیاد وضو ط ہک ے اور جومیٹراور بن ہواے پل 
کرے ورنہ ہے احیاء مو چا ےی :کی کی ایک شل بے ےک ہز جن می ایک یا دہ تی ھکنوا ںبھودرےقذ ان تما صورقوں میں یھنن 
وا وت دی کے لیے اس رت کا احیا درس ت کی ہوگا۔ 

وفی الأخیر الخ فرباتے ہی ںکصورت مل می وک ر کی کی بیا نک یکی ہیں ان یس ےآ غر یل یش کواں 


7 ہے بدھہ لی لا کی کک تل ساد ما 


کھورنے کے علق حدریث وارد ہو ہے چنا عد یٹ شری فک ون ہے ”من حفر من بئر ذراعا فھو متحجر“ ی کی 
نے ایک ڈرا نوا ںجھوداد ہر سے ال سےمعلوم ہوتا ک ہگ کل صرف اا کے اتی خا ننس ہے ک کی ونیبرہ سے 
بھی کی رکا جوت اود روغ ہوجاۓ کاب کین اس حدیٹ تاق علاۓ می نی نکی رائے ابی یں ہے چنا لمددایہ مس ہے 
لاوجودله فی شی من کتب الحدیثء ای رب علام زی ےکسا ے هذا الحدیث مارأيته ولاأعرفه ولم أر من 
ذکرہ ن نہ ا ے میس ےکس وکیا ہے ہاسے جات ہوں اور تی کی ای ےآ و یکو دیکھا ےل نے اس عد ی ٹکو ہیا نکیا 
کے 

1 ر پر ت کے رور ریدو و 9 َ2 کے رو رت 

ولو کربھا وَسَفَامَا لَعَنْ محمد مل لی ان و انه ایا ولو فَعَل اَحَدَهَمَا يون تحجیرا ولو حَفَر اَنهَارَمَا لم 

سق تحجیرا وَإِنْ گان سَقَھَا مع حفر انار گان إ َِیَاءٗ لو جود الْفْعلیْنء وَلَوْحَوطها أوْسَمَه 

بحَيْت يَعُصم المَاء يكن احياءء نه من جُملَة الْتَاءء ودا إذّا برها . 


تتجد: اور اکر ای نے زی کو جورت دی اورسرا بکردیا ت2 امام مٹیا سے مروگ س کہ یےاحیاء ہے او راگ ان ٹیل سے یک 
کا کیا تو یر ہوگیء اور ا ںو کر ا بی سکیا ت کی یر ہدگی اور اگ :امیا ںھودرنے کے ساتھ 
.اھ زم نکی میتی بھی کر دی تو اضیاء ہوگا کیرک پل موجود ہیں او راک ا کی چہارد یوار یکرادکی یا ا پہ بند ہناد یا ئل طر کے 
پالی سے تات ہوجاے و احاءہوگاءکیوکلہ بیقر ےم میس ہے اورابیے بی جب اس مس ڈال دیا۔ 
اللَقَات: 
کربھا) اس میں ال وٹیرہ چلوادیا سس ھت _ احفر یی کھووا ۔ فحوطہاپ اس کےگرد 

دلوار گا ری یعصم چ زک جائے۔ فإبذرھا ای مل ڈال دیا۔ 
”حا کل ے ہابت ہو جات گا: 

صورت ستل ےس ےک اکر کیت نے ار موا کو جوم کر ا کی جیا یکر وی ت ما مم بیو سے مروگ ردایت کے 
مطا نی یکل احیاہ ہوا ین اگرصرف جیتائ یکیایا صرف سم یکی او احا ء یں ہوگا * کر ہوگیءاسی طرب اکر زم نکی نالیاں 
کھورمیں اور ا کی کنیا یہ ںکی تو کی رھ اکر نافیا ںھودنے کے ترس تسای کک کروی ت اب بل احیاء ہوگاء 
کک اب دول طز کک کی جیار ولوار یکروک یا ای رمشو بد ارک اوراے اتاپ کردا نو 
زین پا س ےکفوط موی تو یھی احیاء ہوگا کرت کیا رت اور رکا ا م احیاء سے اور چبارد لوا ری متا ا بن منانا تھی ناء کے در سے یل 
ہے اور چونکہ یتاء احیاء ہے ازا ارد لوار یکر نا او رکرا نی احیا موا 


ip ¢‏ 
ت و 
' قال وَلَایَجورإِخُیا 


E 9س‎ 


خياءِ مَا قرب ب من العام ويغرك رع هل الْقَریَة وَمَطرَحًا لِعَصَادِهم لتق عَاجَيهِمْ 


0 ال و 0ا ا لاک پا سس لا بس ما 


الَا حَقَيقتها أو دَِیْلھا على مابساه فَلایَکُونُ ماتا علي حَقهھمْ بها َة الريي وَالنّهْرٍء رَعَلٰی هذا لرا 
يجوز أن يفطم الامام مالاغتی بالْمُسْلِمیْنَ عَنه كالْملح والأبار ایی يَستقى الاس مِنَهَالِمَا درا ' 
تڑچچه: پاتے ہی ںک جوز م۲ آ اوی ے تریب ہو ا لکااحیاء ہا یں ے بک ا ےکی والو ںکی چراگاہ کے طور ہچھوڑدیا 
جاۓ اورا کیک ہوئیکھیتوں کے ڈالے کے سل وڈ دیا جائۓ :اس ل ہکا کی طرف اا یری ےکی اجس ای یا یل ماجت 
ےن ہے جیا کم جیا نکر سے ہیں پا موا ت نی ہہوگی اس سل ہک راست اوخ کی ط ررح اس سےبھی ال قر ییک حن تلت , 
ہےءای لی را 09-0 کرام کے لیے اس یکو جامگی جانا ہیں جس سے مسلمانو نکو بے ا زک نہ ہو کے 
مک کےکان ادرو وکت ور :جن سے لوگ سی رالپی ماک لکرتے ہیں اس رک لکی دجہے جوہم کک گے ہیں۔ 
اللَاتُ: 
وإعامر پآ بد مرعی پ24 اگاہ۔ ظمطر وو بت طریق چ رات 

غنی پچ بے پہوای۔ وإ ملح مک( آبار واعد بئر ءکنویں۔ 
۱ آ بادگی کے قر بک ز می کا احیاء: 

ورت ستل يہ س کہ وہ ز ین جو تی او رآبادی ے قریب موا یکا اجیاء چا یں سے بک ا سے سانو ںکی مضفعت اور 
ت کی خاطر چراگاہ یاکھلیان وغیرہ کے طود پربچھوڑدیا جانا چا سے کیوکمہ ان دوفدں چیزوں سے ا نکی ضرور ت تلق ہے پا تر 
یق ماتا ہو جک امام وٹ تقیقت حا تکا اتتا رک ے ہیں یا دل ہاج تلق ہو جیا کے ابام ابو یف وی 
تر بآ ہاو یکا ابا رک کے ہیں لپا ےن موات یں موی اور دی ا سکااحیاء موسا سے اک ط رع ےکور وز می کا کی ایا یل 
کوک اس ےکی لان ںی کن شقن ہوم ے۔ 

ای لیے مرا ات مشا کافیصلہ یہ ےکراماما a‏ کےکانء پان ےک و یں اور سای دار مقا مات وخ 1:7 
کے لیے ایی بنا اود ایر کے طور پرد ینا ہا نکیل ہے؛ ای کان چیزوں ےکی مسلرافو ںکی ضرورت ابس رک ہے اود ہر 
ووەچرںش سےمسلمانو ںکی ضرورت دالس ر ہے ا کا ا حا اور اتا درس تال ہے۔ 


م ےی ر الس س۔ 2 4 Ped‏ ےد 2 9٤‏ س2 
َال مَنْ خَفر بئرا فی برب ۾ قله حَرِيْمُهَا متاه اڏا حَفَر في اض مَوَاتِ اذ ن الإمام عنده او باذنه اوبغیرِ 


نہ عَنلَمُمَاء لا 0 ن حفر البيرا اء 


رچه: فرراتے ہی ںکرجنس کی جل می ںکنوا ںکھودا ت کنوی کا حر یم ای کے لیے ہوگا اور ا کا مطلب ہے س ےک جب 
اٹ موات ٹیل اما مکی اجازت س ےکھوداامام صاحب و کے بیہاں ء اور صا کی یکا کے ا 
گنوا ںون احیاء ے۔ 


7 آنْا با جلر(م) 2 ACL‏ ر کک Rf‏ 
الات : 

طحفرپہکھودا۔ وایدر پکنواں۔ و بریةہ جشلء یابان۔ اریم 4 اراکردی مگ 
کڑوا ںکھوونۓے ےت مم ای حلیت: 

گل بارت سے بے بے بات ذ ہن میں رسک ےکور ںکا رکم اس کے اروگرددہ تچ ہکہلا تی ے جوکنویں کےمقوق ماح 
سے تلق ہواور 7ھ دی کے لیےکنوا ںکھورت حرام ہوتا ہے اک لیے ا لکوتم کے ہیں :ور ستل یہ ےک 
اگ ینس نے ار موات میس کوٹ یکنوا ںکھودا تو ا کا جر مکی اس یکھودنے وا کو کا ین امام عم میٹ کے یہاں شرط بے 
بک فراما ما ا O EOE O Se‏ 
مم مل ےکی وچے ے ںک۲وا ںتھورنا موا تکا احیاء ے اور احیاءسبب ملگ ا چ وکھور گا وی ای ز نکا ما کک موا اور 
جب بو ری ز نکا ما کک ہوگا ‏ کمک کی ما نک ہوک 


ال فَانْ گان لعٍ فَحرِيمها ارعن راع لول الغا مَنْ حَفَرَبِیْرا قله ما حول ارعن راع 
ہدہے ورو دو E‏ 


عطا تاي مونل از کل رپ ولع ين ل وپ فی ری وة 
وَل الْمَاءُ الى مَاحفِر دوْتهاء وَإِنْ انت للناضح ََرِيْمُهَا ستو ذراعا وَهذا عندَهماء عند أب 


۱ 
م 3 | کو وو و 


حنیفة ری اربَعونَ ذرَاعًا. 
تن جن :نات کک LS‏ ءال ےک ہآ پ اکا ارش ادگ رای 
۱ ےی ےا ان کے و ا ن ا نے ی ر 
E E DS‏ ےت رض عیسو شید 
طرف لوٹ جات ےگ جواای ےگ مکھود ڈیا وک اورا کرکنواںہینچائی کے لے ہوا اکا م ساٹھ راع ے اور ہے حرا اتان 
یا تا کے بیہاں سے اور ابام ا ویفہ لٹ کے یہاں چالیس ذراع ے۔ 
اللات : 

لإعطن) جانورو ںاہ پل چا لماشیة 4 چ ہاے۔ ار حوۃپچہ:رگی ۔ طذناضح 4 لز منک سیرالی۔ 


9 روہ 7 ماجہ عن عبداللہ بن مغقل رضی اللہ عنہ فی سننہ ۸۳۱/۲ برقم .۲٤۸٦‏ 
کنو کا رکم کیا ہوا ے 
تمعن او زط رک 2ے کے اح و ہکنواں چومویئیوں اور انورو ںاو پال پلانے کے لیے نایا جائے اض ح وءکنواں 


(SIL و یھو ہے پ ہد سا‎ ei 
ہیی کی یرای کے سل مووا اور بنایا جاۓ مورت ستل ہے ےک ہاگ رکنواں جانورو کو بای پلانے کے لیے موو ا ں کا م‎ 
چا یں ذراغ ہوگا کور حد بی پاک مل ے من حفر بئرا مما:حولھا أربعون ذراعا عطنا لماشیتہء “اگ چانو رو ںو‎ 
ا پلانے کے لی ےکنوا ںبھودا جا ۓ و ا کا جریم لاس ذراع ہوگا اب یہ ھا یں ذرا غکس طرف سے ہوگا؟ اس شس اختلاف‎ 
ہے ایک قول یہ ےک جموی طور پر پال ذ راغ ہوگا لیکن پچ قول بی ےک ہر ہرجائب سے مالس مالس ذ راغ ہوگا کیہ گرا‎ 
ےکم ری ہوگا ق یک کےکنو یں ک پان دوسرے کےکنو میں میں رای کر جات ےگا ای ل ےک لن نم موی سے اورقلست ذ را کی‎ 
مورت بل پان کے رای کر ےکا قو کی اند ایشرد ہنا ہے اکا لیے ہر طرف سے چا ینس ذ راع مر یی شی نکیا جانا یتر ے۔‎ 

وان کانت الخ رہ سے ہی ںک ہاگ رکنوا ںی کی میفیائی اورسرالی کے لیےکھوداجاتۓفذ قرات صا نین مہا کے ہاں 
ا کا کم ساٹ ذ رام موگاء اور امام کم مٹیا کے بیہاں اک کم پا ی ذ راغ ہوگا۔ 
لها قو ° اق حربُم الي َمْس ما راع وَحَريُم بير لعن رون ذراعا حربُم ر الاح 
عون رعا وَل حا الله إلى أن َير 5ا ِلاسیقاء وقد يطول رکم وبر القن لاسء من 
تنم : رات یں پچ کی رم لآ پ کا پارشادکرابی ےک ےکا مرک بای سط(٭۵۰) ذراع ےہ عط ن کم 
جا یں زرا وھ" ا کا رکم ساٹھ ڈ راغ ہے اور ای لی ہک اس یس بھی بھی سیرالی کے لیے چو پا کو چلانے کی ضرورت 
پڑنی سے اورری کی بی ہوجائی ے اود ےک باتھ سے پان پلانے کے لیے ہے اس لے ماج تکم ہ گی اپا ناوت ضرور ات 
اللغاتث: 

مإعین پش ابی کواں۔ [عطن ) جاندرولکو پالی پا ناض ح € م۲ نکی رال ایسیر ی لآ سے ۔ 
ظرمغاء 4ری _ 
0 اخرجہ ابوداؤد فی مراسیلہ۔ 
صا نکی و گل: 

تفرات صا ہین یڑ کے یہاں یراک 3 اھ ڈراغ سے اورای پر پ ڑکا بیارشادگرا ی نل ےکن ےکا 
مر پاچ سو(۵۰۰) ذراع سےہ پ عفن کا پا کی ذداغ سے اور ہیر نا کا رکم اھ ذ راخ ےہ اس صد یٹ سے ا نکی وج 
ادلا ل ا رح س کرای می وا ع طور یہنا کے لیے سا شھ ذ راغ تر کیا گیا ہے لہا ہم ن بھی ہنا کے لے اھ داع 
مقر رکر وء ا سے کی ناد رر ی نی کےا کی بن نے اؤ زی ھی لی وہای ےاور 
ظاہر ےکہ جب ماھ ذ راع حر ےکا و تھ ر ایی ط ررح ال ہو چا ےکا ای لے ہیر ت کا رکم سا کے ذ را بھی ہوگاء ای 


(EEE سج جچ ھکر‎ SSIES aig 
کے مرخلاف بی من ںات سے ڈول کہ پا پلایا جانا ہے اراس میس چو پا یہد چلان ےکی ضردر تبھ نکی وی ء لایس‎ 
یس ماج تم ہوگی اس لیے ا کا یم انس ذ رام ہوگا اک یکن اور بی نام می فرقی وا ہوجائۓے۔‎ 


وله ما رامن َر َء العام الم لی قله العمل به لی عِندة بن حاص امحل في فلم 
العمل یہ ون الاس بای اِسِْحْقاق الْحریمء ی عَمَله فی مَوْصِع الْعفْر وَلاسِْحْقَاقِ بهء يما الَكَقَ 
عَليه الْحَدِيكان رتاه وفيا تَعَارَصّا فيه حفطتاة وت قذ قى ِن الع باضخ ومن بير الاح 
بل مُت احج فيوما وَيمُكة ابر لر حول ار ايحا ج إلى زياكة مَسَاةٍ. 
تنجد: اورامام الونیقے وای کی دل دہ عد یٹ ہے سے ہم روای تک کے (اور ہے صد یت ) لف سی فعیل کے ے۔ اوروو عام 
نس کےقجو لک نے پراورجشس کے پراتھاق موا نشم ریز کے بیہاں اس خا می سے بتر سے جن کی تیو لیت ٹیل اور 
پر لکرنے میں اختلاف ہو اور ای کک یک تیا س میم کے ا خختقاقی سے ماع ےکی کھودنے وا ےکک لکھودن ےکی چ یس 
ہے اود ا نات یکل ب یکی وج ے ہہوتا ےاپزا چس مقدار می دوفوں میں فن ہیں (وہاں ) ہم نے تیا سکوتر کروی اور 
مقرار یں دونوں مرستیں پام تارتل ہیں دہاں ہم نے قا یک رکفو رکھا سے اوراس نی ےکی ہیر سے اونٹف کے ف راہ بای 
ل جات ہے اوی ہینات سے پات کے ذر بیج پان الا چاج لپزادولوں شل حاجت برابر ے اور اون فکوکنومیں کے ا روک رگا 
کن ہے اس لیے زیاد سان تک عاج اش ہے۔ 
اللات: 

فصل )یل اضاذ ودای 4ا نارکرت تالف ہے۔ حفر کودت۔ یدیز 64ے طبعیر بی اونف۔ 

ام صاح بک دمیل: 

۱ یہاں سے امم بی کی وکل جیا ن کی کک حاص٥ل‏ یہ ےک۔امام امم وای کی دی لآ پٹ کا اش کرای 
ے من حفر بئرا فله مماحوله أربعون ذراعا ن جس ےکتوا ںکھودا ال کے لیے اس کے اردگرد ایس ذ راع ہے اس 
حربیث سے ابا ممم وی کی دجہا ند لال اس طود پہ ہ کرای کے اروگ روکھورنے وا نے کے لیے مطلق لیٹس ذ راع کم مقرررکیا 
گیا ے اور یرن ادر چ ‏ نات کیکوئی تی میں ہے بلکہ یم عام ہے اوق علیہ سے او رحط رات صا ین بی کی یی کرره 
عد یٹ نای ہے اوزاف فیہ ہے اکن لیے اس ردایت کے مقا بے یس امام کم ولیہ کی ردای تکوتر بی موی کیو ابا مم وھ 
ک ضارط ہے س کہ دہ مام جن کی تبوایت ہاور پک لکرنے راان تووم اف لتول ومول 9 اورا yr‏ 
ےہ اس لیے 1 و بے اتان ینز رٹل ۴ت ہے اس لیے از رویۓ تا جریم کا اختراقی ی یں ہوم جات یون 
کٹا ںکھورنۓے وا ےکا کل رشح عفر ہوجاے اپا ا سکااضقا بھی مومع ریک کر ودر ےا 091 پک می رک کا 
اتان مب تکیا گیا ے اور ىا خقاق ایس اورسانٹھ ذ راغ کے بایان دا ے لپنراچہاں مقدار سے میں حدیشیں تفن ہیں 


3 ایا برض ھتہ R (ETS BERA‏ 
ات ہم نے تیا کو کر دیا سے اور چکگ پاک زرا یں اعا دی تفن ہیں اس لیے پال ذراغ رکو یک ر عقر ریا 
ہا ےگ اور چہاں اعاد یٹ تتش اور تیا رش ہیں وہاں جم تیاس پک لک میں کے اور چوک سا کے ذ راع ےس یس اعادیت با ہم 
توا رش ہیں اس لییے دہاں تیاس پک لک میں کے اوسا کے ذ راع کم کا جوت کی ہوا 

وومر ی شی دل یہ ہےکہت ری مک یاقلت وکشر تک داردمدار عاجش تک قلت وکثزت پر سے اور یہاں سن بی کر اور بی ت٤‏ 
کی حاجشت بداب ہے ؛کیوکیہ ہنا نج سے پات کے ذ رجہ ف ال جانا سے اوریھی بی عطن سے اونٹف کے فر لہ پان کی ای موف ہے 
ال ے چب ا ران ماء کے وا لے ے دولوں یں صماوات ےلو مقار رم کے جوا نے ےکی رروں شع ادا گی اوررولوں 
کا پاک ذ راع ہوگاء اور چا سگ ڑم وا کنو یں کے ار کروی اون ینھکر پا فی یتاکن ہے اس س کت ذراع اور 
کم اف تک اضر درک مان ہی 


م دل7۔ 


ا ٌ2 کو ص سے ای ۔۔ مھ بب - 1 سے کک خر 
ل ون گات يا ريمه حمس هة راع ما روء ون الَاجَة فيه إلى رياكة مَسَاقٍَ ن لعن 


تخر ج لارا قلا بُ من مع يجري فيه مء وَِنْ حَوض مَحْمَعٌ فيه المَاء ومن مَوْضِع يَحْری فيه 
الى الْزَرَاغَةء فِلهٰذا مدر بالزِيَامَقِء ر رالتقدير تا مان با بالوقیْفء راصح 0 حمس مالّة فراع هن ت3 
جاب لِمَا رتا فى العَطنء ء رالذراع هو ال سرَة وقد باه من قبل » وقيل إن التفدِيْر فى اَی وَالیْر بم 
ذکوناه فی أراضيهم لصَلابَة بهاء وفى اراضینا رخارة فيز داد كى لایتخول الماء إلى الانى فیتعطل الذرل. 
تزچه: فرماتے ہی ںک اگ رکوکی چش موتو ا کا جریم پا سو(۵۰۰)ذ راع ہے اک صد ٹک وجے جو ہم روای کر گے ء اور 
ای سے کہ ای میں زیادہ مساف تک ضرورت ےہ اس ل ےک چشمہ زراعت کے لیے کال جانا ے ہڈا ایک ایی چک کا ہونا 
رور ےک یں 0 کہ اور ایک جو ش کا ہوا روری ےک میں ن م ہو کے اور ایک اورچ کا مو رور ےنس سل ہو 
کہ نکی کی طرف سک ای لے ا کو یار کے ساتحمقد کیا گیا ے اور پا سو(۵۰۰) ذرا مکی تمیق فی ہے اورا ہے 
س کہ جرطرف سے بے پا سوذ راع سے جج اک ہکن اق ہم بیا نکر کے مہیںء اور ز راوہت رہ ے جے ہم اس سے ییا 
با نکر کے ہیں اور ایک قول ہے ےک کے او رکنو میں کے تحلق مما ری بیا نکر وہ تق رب ابی عر بکی زمینوں ہے تلق ہے یر ان 
شی موی جک جا تی ار ول ا لان ذاش ہا در ےکورف پل د داد ۱ 
ا پر ۱ 
اللَات: 

طاحین 4 چشہ۔ پذیجری یہ چت ہو تو قیف شار کا جا فی ی تی د ہونا۔ طاصلابت ن فار خاو ةز _ 


0 ا جیما جال ےڈ (LOTSA BEG‏ ( 
ےک م: 

مورت مستلہ ہے س ہک اکر کیت نے پانی کا چش کھودا تق اک یم پان سو(۵۰۰) ذ دا موک کیرک صد یٹ پاک می 
ے حریم العین حمس مائة ذراع ن چٹ ےکا مرن باج ۵۰۰(۶) ذراع ہے کے کے حر مکی مقدار کے ج و(۵۰۰) 
۳ ر ا بکی جا ہےاہرااس کے لے ز دہ مکی ضردرت ہوگی اک بای کے بے 
ال کے ںی ہونے اوی ہونے کے بعد ایک چک سے دوسرکی چک ن تت کی طرف کے کے مقامات بنائے چا یں اور ے ور گام 
اپنے تم میس انام دیا جاۓ اور ظا ہر س کان امو رکی انام دی ای وتان ہوگی جب ےکا مھ مم زیادہ مو ای ے ہم نے 
ےکا میم پا سوذ را ں تی نکی ہے اور نی ن بھی تو ئی ےی شع تک ہاب سے مق رکردہ ہے اورعد یٹ باک سے امت 
ہے اوک طط رع مم ن کا می بر چہار ہاب سے چا کی ذا ہے ای طرں ا تقو کے مطابقی مرن نبھی جرطرف ے با 
ا ذراحڑے۔ 

والذراغ هو المكسرة الخ فرماتے ہی کڈ را کک روک و کے ہیس جن ں کی سیل ہے ےک عرب میں ددم کے ڈراغ 

تھے 

)۱( ذدا کر پا کک س کے وغیرہ ناپ جاتے تے۔ 

(۲) ذراع ساح ت جس سے ز ان وی رہکی پش ہون یھی اور فان کرام کےکلام میس ججہاں ذ را کا یا سے وہاں 
اک ےگ وذ را کال ہی مراد ہوا ے اورا یکوکس روگ کہا چات ے بے را یٹ ی یا چوٹیں ( ٣٣‏ ) انیو ں کا ہوتا ے اور 
آ کل کے حاب سے ا لک قد ارتم فکز سن انار (۱۸) اچ ے۔ 

وقیل إن الخ فرات ہی کن اور یر کے تاق رک کی جومتقدار ذرکور سے وہ اہی عر بکی زین ے تاق وتان 
کی زیت موی یں اور پا سو(۵۰۰) زرا کیام سے پان فوط مہا تھا اس کے برضلا ف ہمارے علاقہکی ز ین ( ن 
ینان وہر ہ کی ز ین ) چوک رم ہوٹی ے اور ایک ل سے دو ری کی زین کک پال کے نے اور رت کا تو کی اند یش ہتا ے ال 
ےنرم زمینوں یں تی مکی قدا ذ راغ سے زیادہ ویک ای کآدٹ یکا پان دوسر ےک زان اور اس کےکحیت شش نہ جائے اور 
یکرو بے نال رہن نمو 


قال فَمَن اراد أن حفر فی ئوقا مع گیل إِلی تفوت حقو وال یہ هدار احفر 
ملك ریم صَرزْرَة تِن لقاع بوس قير أن صرت فن بلكه. 
ترچه: فا ہی ںکہ جو کنو یں سے کم کن ںکودنا چاچ اسے ال انٴل سے ردکا سے گا تاکہ یہ پیل کے لواو 
ا ا نل رف سح یت ر کے پش لکنا ںکھودن ےکی وجہ ےریم کائبھی ما تک ہوکیا سے 


اس سی ہک اسے اس 7کم سے فائدہ عاص یکر ےکی رت ضروری ےء لیا دوس رخ ضکوا کی یک میں تصرف کا اغتار 
کی ہوگا_ 


و ناب رم DIN‏ تی با (EE OTS‏ 
اللغأث: 
فإیحفر ود ے۔ فإتفویت لورت لرا ۔ خلال غل ڈالتا_ 
کس یکی رکم میں دوس اکنوا ںکھودنا: 
صورت ستل ہے س ےک ز یلد نے ار موات می سکنوا ںکھودا ہے نے تلا ہر کو کو بی کے سا تج اتی اس کے حر کا بھی 

الک ہوگا کیونک ریم کے بخ کنو ہیں ہے اتنا وہ ٹن ہے ادا میم کا ا کک مون حفر بی مکی ضرورت ٹیل سے ے اب جب زیر 
کنو یں اورحریم دونو کا ما کک ہے و پچ ریک کے لے اا حر کم میں دوس اکنوا ںکھوونا ہا یں سے اور اکر وہ اس طرع کی کم تکرتا 
ہو اسے اس سے باز رکھا جات ۓگ »یوگ ای اکر نے سے یکل حاف ر یں ز ی رکا ن فوت ہوگا او رکو ی سے استتفادوہکمر نے میں اسے 
غل اور رح ہوگا اس یب رکوا یکی کیت مم تر یکر نے سے رہکا چا ۓگاءادر پھر التصرف فی ملك الغیر باط کی 
ضا شی ا لک اعت بی کااعلا نکرپ ے۔ 


e 1‏ دو را رس ے۔ < تج دی 7 ورد 2 2د 2f.‏ ود وہ 
گان احفر حر ير في حَڏ حربُم الاولی لرل أن يصح تبه ترما وو راد خد انى في قل 
ئه ُن ياخدَه يسه ن راه جتاية حَفرہ ما في الكتاسَة بها في دار عو فَإلَه بُْحَ برفيهاء رَقِبْلَ 
رم ۔ رن فو رپ ر 7 ۹۹۹ھ ا و ےر ب ورل وو ہے و 5ے 7 
يَضَمَنةً النقَضَان ٹم يكبب بنفےه کم اذا هدم جدار غیرہء هذا هھوالصحیحء دَكرَهُ فی أدب القاضی 
و ارہ کے سو ر پ9 کی ر 
لِلصّافِ مييه ود كر ريق مَعقَة النقضان. 
زچه: راگ رکسی دوسرے نے پیکنومیں کے جریم می ںکنوا کھووا ت سکن سکو ران س ک روہ از اتر اسے پاٹ دے اور 
اکر وہ ای لیل می دوسرے سے مواخذ دک رن پا ےت ہیا سب کہ لے عاف رکواا ی با تک ت اکل س ےک دہ دوصسر ےش کو پاٹۓ 
کے لیے ماخ کر سے اس لی ےکہاس کے گھودنے کے جر کا ازا بھی ای سے ہوگا اہی ےکوڑے مم :وتا ے جب اس ےکوئی 
۲ ھ0 یس ڈال دے و ڈالیے وا ےکواس کے اٹھانے میں ماخو کیا جات ۓےگاء اور ووسر تول ىہ ےک دوسرے مار سے 
ضا نکا ان لے نے پل رازخوداسے پاٹ دے کے اگ رکو دوسر ےکی 7+ ے امام خصاف نے اسے ادب 
اتکی یں بیا نکیا ےا رنقصان ہنی ےکا میمش میا نکیا ے۔ 
اللَات: ۱ 
لإ احتفر کدرا تبر ع لامعاو الکناسة ڑا ڈیو خذ پگ رف تک جا ےکی ہد چاو رک مگرادگی_ 
دور ےو کو ما ٹ کی ڈمدارگی: 
اف 2یسی ا و 

صورت ستل ہے س ےک اگ رس یخس ےکی ےکنوی کی ریم یں دوس کتوا ںکھوددیا و ان سے بس ہکنوی کا جو ما نک ہو 
اسے چا کہ جات یت کے ڈرو معاطرن و کرد سے اورووصر ےکا ورا ہو اکنواں ئل پ لکر پاٹ نے بیشن اکر و وما لت 


2 آ ناب بل ےا کرت رک ا یا ترز میں یآ ارک ام 
اوراحان ب راک نہ ہواوردوسرے خا کرای کے سی ےکا طزہ ھائ کے لیے تیار موتو پچ راس سے میس دوقول ہیں_ 

ا پہلاقولل بی ےک وہ ووسر ےت سے ی ا یکنو کو ےکا مطال کر ے »کوک ج بکنواں اک ن ےکھودا ےت ا یکو 
پاٹ کا کا مکی وی انام د ےگا ییے اگ رکو یئ شکی ےک می ںکوڑ اک ہک پیک د ےلو ہے وانے پر کی دوکوڑااٹھیانے اور 
صا فک ر نے ےکاد ہا ہوگاء ای ط رح صو رر سیل بی لچھی جس ےکنوا ںٹھووا ہے وی اک پا ےکا کی ۔ 

۴۔ الیل میس دوس راقول ہے ےک افر اول حاف رٹاٹی سے اپے نک وی کے نتصا کا ان نے ےک سورت ہے موی 
کد ورا نوا ںکھود نے سے پل اور بع یش ا کی تمت میں جوذرق ہو وہ اس ے وصو لکر نے شا دوس اکنوا ںکھورے چانے 
سے پیل اکر پیل کنو کی ہے رت E‏ ت ڈ راھ سددہ چا ےلو اب عافراول دوسرے ماقم 

سے پا کی دد پیک مان نے نے اور پچ رازخوداں کےکھورے ہو ۓےکنو ی کو پاٹ دے کے اگ رکون شس یکی دلوا رگرار ےا 
70 ٰ َو وانے سے ا کا 0 ص ئ) 020 
بھی افر اول ماران سے ان کا زخو رکو کو پاٹ دے۔ 

او کک ہے اورامام خصاف نے اسے اپٹ کاب ادب القاصی“ 
ٹیش جیا نکیا ے اورا یکناب میں انھوں نے نقصا نکی شناخت اوران لی کا کور وط ریق کی یا نکیا ے۔ 


و 7 ان 7 1ب2 ہگ بدو وہے 
۱ ¢ 


عَطبَ في لی فلاضْمَانَ فيه _لانه غير هتعد ان گان ادن امام تگاهرء وگدا إن گان بغیراذنه 


سے م53 دو ے 7ے 


متته راز ای عتا ا ر لعطر: تحجیرا وهو مو سیل تة راذن الا مام وما مَا كانَ 
امه بدونه وَمَاعَطبَ في الكانية فيه الضَمَانُء ان حَیْثٗ حفر فی ملك غَیرہ. 

تتجد: اور مسل کنو یں مکو چز پاک ہوجاے تو ای میں ضا ن نیس ہے کیرک مار اول زیاد کہ نے دالا او داگ یز 

اما مکی اجازت سے ہو اہر سے اور ایے تی اکر اما مکی اجازت کے لغ رہوحعخرات صا کین با کے ییہاں ء اور امام ایز 

یہ گیا طرف سے عذر بی ےک وو رر ترارد نے ہیں اوراما مکی اہاژزت کے رز ات پر ہے اگ چرعافراجازتامام 

کے بی ران لک ما لن کی بہوگاء اور دوسر ےکوی یس جو نز پلاک ہوجاۓ اس میس مان واجب ہے ٤کیوکہ‏ دوسرا ماف راس میں ظا م 

ہے انس ب کرای نے دو سر ےکی میک یں توا ںٹھورا ے۔ 


للَاٹت: 

لإعطب ) پلاک ہوگیا۔ احفر پہکھودن ہکنواں بنانا ولاتتحجیر اہن لصو سکرناءنشان زدہکرنا۔ طامتعڈی 4 
تیا م جرو ر سےتاو زک ے والا۔ 
زور ہ پا اکووں :و کی کےگ رک رص رجا جا ےکا متلہ: 


ساب ا یں ان حور ےت ات ا اک نک ا 


و آٹاصلم ILS AER SDSS:‏ و 
جانور وخر ہک کہ ہلاگ وچا ےو ای کون ضما نہیں واجب ہوک وکر ا یکنو سس کےکھووتے یس عاف راو لکاکوئی جر میں سے 
ای سل ہک ال نے ای موات شل ےکا م انمجام دیا ےڈا وہ ا۴٠‏ کک ہے اوراپنی لیت می سکنوا لکھودنا جر میں سے ءلیقر اس 
کی ک ےکر نے اورمرنے سے ما نی واج بک ہوک صا حب پرای غر ماے می ںک عم دجو ب مضا کا ما بل ای وق ا ہراور 
نار سے جب حاف رادل نے اما مکی اجازت س ےکتوا ںکھودا ہو کی کرای نے اما مکی چا زت کے بغی رکنوا ںکھووا تی تو حطر ات 
سا شان ج ےہا کے بیہاں ا صورت می بھی اس پرضما نیش جوگاء ای س ہکا ن ہزات کے یہاں موات کے احیاء کے لی ازن 
امام شر یں ہے ملین امام تفم وٹین کے یہاں اھیاۓے موات کے لیے اذ امام شرط ہے اس لیے ان کے بیہاں تو ای مان 
٠‏ اجب موتا چا سے ین امام نشم ولیک یہا ںبھی اس پرعوان نی ہوگا اس سل ےک امام انلم وی فرش یکنوا ںکھو نٹ ےکواحیاء 
نہیں بتر قراو نے ہیں اور امام کی اجازت احیاء کے لیے شرط ے کر کے لے چنا نجرام مکی اجازت کے یرجھ یمر 
چا اور درست ےء ہڈا جب ا ےگ یاد بول عافر کے لے درست ےل کنوا ںکھور نے بی و وسور یڑ ہوا اور جب 
تح ری کیں ہوا تو ال انی یں واجب ہوگا_ 
وما عطب فی الغانیة الخ الىك مال یے س کاک دوسر ےکنو می می لگ رک رکوئی نز ہلاک مو چان ہے نو دوسرۓ عافر ر 
ان داجب ہوگا ءکیوکلہ دوسراحاف را سرت یی رم اورمتتع رک ہے اور ا کا سب سے بڑاجرم میا ہ کرای نے دوسرے کے ریم اور 
ا کی ککیت ‏ کا ںکھودا ہے۔ 


ون حفر اَی برا وَرَآءَ ریم الولی َب ماء ار اول لشَیٰءَ عَليءِلَه عير من فی عَفرقاء 
٠‏ وللثانى الَْرِیمٌ من الْجَوَايب العلائة ذُوْن الاب الول سب يك الافر الول فلہ۔ 

تنجد: وراک یکنو یں کے یم کے یی دوسر ےی نے کنوا ںکھودا اور پھر یکنو کا پانی ٹم ہوکیا ت عاف رما نی برکوئی 
نما نیس ہوگاء ال ل ےک ہکنوا کو نے میس دہش نیس سے اوردوسرے ما کو پل چا بک وچو کر بقیہ ہاب سے جریم ےک 
وتک پیل ہکنارے میس افر اد نکی ایت قد م ے۔ ۱ 
اللات: : 

! غحافر کو رۓ دالا۔ زر اء) چیہ پل ہونا۔ 

دو اکنوا ںکھودنے سے کس ےکا انی خنک ہو ہا ےکم : 

مورت ستل یہ ہ ےک ہاگ رک یٹس نے پیل افر سےکنو میں کےت ریم سے اک اود باہردوس کنوا ںکھووالیکن اس ووصر ےکوی 
کک کحھدائی سے پیا ہکنویک پان ی سوک ھکر تم ہوکیاتذ اب دوسرے ماف کو ضا نک واجب ہوک گرگ جب دوسرے عافرے ماف ' 
اول کے۶ یم سے باب توا ودا و اس ن ےکوی دی کی اور جب ال کی طرف سے تحایس پا یکی ق راس برا نگیو ںکر 
داجب ہوگاء را ستل پال ےش ہوک ت ہے می ادرانددولی چیہ ہے اوراس می عافرٹالی کاو یل ل نیس ےہ اس لے ای پر 


رر O Hi‏ ک کل (LTS AER‏ 
ان واجب ہو ےکا سوال یٹیل پیړا :وتا الہ اس افر ٹا نی کا ےم ہوگا و صرف تن طرف سے ہوگا پو طرف سے جو یہ 
کنوی کی رم سے صعمل موا ی طرف سے اسک بی میں ےگا یوک اس حص کی طرف مافر او لکی کیت مقرم سے اپا ای سے 
ینان سکی جا ۓگیء اور ہے پاک ہے بی ہے جی ےکا نے مارکیٹ م سکیٹ ےکی دوکا نکی اوراس کے ل میں دوسرے 
کک کے کی وکا نکھول دی اور ووسر ےکی دکان زیادہ لی اور بل کی تات يار بی تاب دوسرے دکاندار ول 
ا نک داجب موک »کرت دوتع ر یں ہےء ووتو ایی قم تک کیا کار پا ے اک طرح صورت ست ہیں ماف ہگج یکوئی مان یں 

واب وی > بوک ووتعری یں ات 


کے 7 ہے ے s4‏ | و ور 
2 


رد لاد ا بت تر ر رر درو 6 ال ام پر وا 0 2 یی و 3 اف 
والقناة لها حريم بقدر مايصلحهاء وعد محمد دمي انه بمنزلة البير فی استحقاق الحریم قبل هو 


ا ت 


95 بو 


و و کہ ہا حسم ر مد ھ۶ و د EG‏ ت 72 و 
عِنذَهمًاء وَعندۂ لاحَرِیمَ لھا الم يَظهر المَاءَ على الارضء لانة نهر فى التحقيق يعر بالنهر الظاهرء الوا 
رالْمَاءِعَلّى الب 


3ے و 2 وب 2 ہے عائے ر و 


عند ظهر رض هو ؛ رة فيدر حريمة بخمس مائة ذراع. 
ترنجد: اد رکا ےکا جریم ا مق دار بش ہوگا جو ای کے لے مناسب ہوء اماع مھ واوا سے مرو ےک اتات کم می ںار یز 
کنو ی کی ط رع ہہ ایک ل ہے ےک ےسا ین ےٹناک یہاں سے اور اماما کم وای کے میہاں ج بکک فی ز کن راہ رنہ ہو 
ال وش تکک ا سے تر میں لگا ء اس لی ہک کار بھی درتحیقت ری ہے لپا سے ضرا مر بتاک کیا جا ےگا مشا رک نے فر مایا 
کہ پیا کے ز بین پا ہر ہون ےکیاصورت می کارب جو مارنے وا لے کے کے در سے میس ہوگا اورا کا م پا سذ راع کے 
ات مر رہوگا_ 
اللغاث: ۱ 
لإقناة) نالیء زبرز کن ٹک »کار طاعین 4 چ فإف و ار ةا کے والاء اٹ نے دالا۔ ڑیقڈر چ انراز ٥کیا‏ ہاے 
گا شر کیا جا ے۴ ۔ 
کار کر 

گل عبات سے پیل ہے بات ذ٢‏ بی رک ےک قا اس مرکو کے ہیں یں کے او پر سے پاا شر چ عاد ا گیا ا 
تچب سے پاٹ د گیا واو راا کا اوی حص کا ہوبصورت ستل ہے ےکپ اورمعتتقول کے مطال کارب اور کواش مقار س 
جریم لگا ی ا سکوضردرت ہوگی اور رست اما مکی صواب دید موقو ف ہوگاءامام ینس مقرارکومناس بک ےگا ا ےتا 3 کے لیے 
کرد ےکا اما موقو سے اس سس بس ایک روات ىہ ےک اتتا کم کے جوانے س ےکا ےکا م ہی رکی طرح سے ابزاج 
کا سے وی ا کابھی ہوگا کان ےسا یں ےتا کا قول ہے ء ودنہ امام عم یٹ اف مان ہے ےکم ج بتک قا 3 ای ظاہر 
نیس ہوگا اس وق تکک اسے مب نیس ےگا کیرک انی اہ رشہ ہو ےکی صورت میس اس سے استتفمادہ الکن ے اور جب تا سے 
اتتفادہگییں ہوگا تو چم راس کے لیے رک مک کی ضرور ت نیس موی تاب میں میا نکردو و لا اگل بد ےک کار بیز ریق نہر 


گے ع5 2 
لة عين فوا 


7 ٴا ہل برق الہ لیے ےہ ےکی یلام ھرزسینو ںکیآپا وکا ریا کے اام @ 
اپا اس ٹم رطام ہق کیا جا ےگا اور کم کی جومقدارض را ہرکی ے تی ا سک یھی ہوگی بش ریہ ا سک پالی ز من طا ہے 

قالوا الخ فرماتے ہیں مشا کی رائے ت ہے ےکا قاۃ کا پان من تاب ہو ہے روہ جل مارتے ہو ہے چنشے 
ےم میس ہوگا اورک ےک ریم پا سو ذ راغ ہے ء لہا ا کا حر مبھی اض ذراغ ہوگا۔ 


ہر کا رگ گار و و کو رز مر ر وق تر ر ہو رط د عو ورد ےر ھے ضر روےر دے ہے 

والشجرة تغرس فی ارض مَوَاتٍ لھا ریم ایضا ختی لم یکن لغیرہ ان یَغرس شجکرا فی خریچھاء انه 

يَحْتَا ج إلى حَریٔم له جد فيه رة ريضعه فيه وهر مقذر بخمسة افْرُع من ل 

ار چھا: اور وہ درشت جوارئِ موات مل لگایا جاۓ ال کے کی کم ہوگا بہا ںک ککہ دوسرے کے لیے اس درشت کے 
ر ٠ ۰ ٠»‏ : 

تم مم درشت لان ےکی اجار ت کیل موی وتک درشت لانے وا ےکو ایک ای ےترم کی ضرورت ہے جس مس و وبکل چا اور 

رک ادر یرم طرف سے پا ذدا] کے ساتحدمقدر ہے :ای کات عد یث وارد ہو سے _ 


اللغاث: 


7 9 27 ررے و دو 
فيه افر جائب: به ورد الحدیث . 
ہے کے ا ١‏ ا 


ورخ ٹک 7م 

وریت متلہ ے سب ھک کی طر حکنوی »کے او رہ رور ہکا کم ہوتا سے اک ط رع اگ کوئی اک اش رات مین رخ 
ےلو ا کا بھی ریم ہک اور ڈور 0202 کے یم میں ورشت E,‏ اک ا A‏ 
یی یم ہو ےک وکل یی ست ہک درخ ت کل شائیس اوھ أ دع یل ہا ہیں او ریکل کے مرم میس ان شاخوں کی لک فک ای چ 
گر تے ہیں اب ئا ہر ےک اکر درخ کا یی مکی ہوگا و ا یکی شاک دوسر ےکی زین یں ہو کی اورا نک یل بھی و ہی سکم رے 
گا جو فتنہوضسادکا سبب بن ےگا اس نیش رات نے ہرددخت کے لیے پر ہار جاب سے با پا ذ دا م قر کیا ے اور ہے 
وق ے عد مث س ےکی خابت ہے چنا چ ابوداؤدش ریف میں جفرت ااوسعیدخدری کی عدیٹ ےک کون ہہ ے ''اخخعصم الی 
ابی فإ رجلان فی حريم نخلة فى حدیث أحدهماامربها فزرعت فوجدت خمسة أذر ع بقضى بذلك“ سحن 
ور کے درت کے م کے تخا روآ وی اپا اسک کی ی خدمت مس نے اس رآ پا نے ا کی پیش کم دیا 
چا چ جب م نے نپا تود ہک پا ذا گلا ءا حدیٹ سےمعلوم واک درخ ت٤‏ یم اذ را ے۔ ٣٣۵/7‏ ) 


و-ودھ 3 9 


ال ومارك ارات اَرِالدَجْلة وَعَدَل عَنه َء وَيَجُوْر ود لہ َم َج حيو إا جة الام إلى کن 
تهر وان گان جور أن َع إل ھر گالموّاتِ دا لم کن حَريْما لامر لس فی بلب اح و 
هر المَاءِ دقع فهر عَيْره هو الوم فى يد الإمَام. 

تنجد: دیا کے رات اور وجل نے ج چ ل چھوڑ ری ہے اودای سے پان کی ہ گی ہین ا یکی طرف نی کا اوش ن وتو 


ر ناسل برق (OLS BERI SPIES:‏ 
ا کا احیاء ہا کیل ہے یوت عام لوگو ںآ وای کے نہ رمو ےکی ضردرت ہے او راگ ای طرف پاٹ کا لو ئن ہو وو وای 
کی ہیی حا رای ہو ای ل کراب کیک کیت می ہے کہ پل کال دوسرے کے لود 

۱ کردیتا ہاور اب تو وہ ابام کے ٹیش مس ہے۔ 


الات : 
لإعدل 4 4ر گیا عو د ہچ وائ لآ ا إعامر 4آ بادکی ڈاقھر غل 
ورال کے مت روک راستو ںکااخیاء: 
سورت ستل ےس کہ ددیاۓ د جل وفرات او رگوئی یڑا درا اگرسی جے او رکنار ےو یموڑ دے اور و ا ں سے ن کی شم 
وچا کے فو ووموات ہوگا یا کی ؟ اورا کا احیا کی جائز سے یں ؟ اس لے ایل بس ےک اکر اس تہ دوبارہ پان کا لوٹ اور 
. ددیا کا ای کوکی مغ تا سن ہے اورا کا احیاء جائ یں ے »یوگ جب وہاں 0 کاو 
کاامکان ہے اہر کرای چک چھ یحم دای ہوگا جودد یا کا سے اور در یا ٹل عامرۃ لین کامی ے؛ ا اس می بھی س کات 
ب اوک نا 1ری کے لے ا کا احیاء انیل ہوگا۔ 
اورا دوس یی کل موسق اس چ لی لوٹ کا کان مو یری داعا جات ےک کہ دہ می یآ باو یک ےم سے ںار 
کی آ باو یکا کم ہوگ تو کی ا کا احیاء ہا یں ہوگا کک اکر وو کہ انی نای مواو ر یآ با و یکا تر ت موتو اس صورت میں ال 
کا احیاء ہا تہ ہوگا ءکیوفہ اب وہ موات کے م ٹیس ہے اور موا کا احیاء چا سے اور اب و کیک لیت یں کس سے اورا سے 
پیل بھی دوس کی کلیت میں نمی تی یرنہ ای سے پپیلہ انی اس ےتالب تھا اور انی کا غلب جرطرع کے تسلطاہ ترف اورخل یکوت 
کرد یا سے ہمعلوم وا یڑا E‏ ا او تن 
کااحیاء جات ے ج بک ترات صا ین اتا کے ہا ںآ اا زت ابی رورت نہیں ے۔ 


ل ومن کان ههر فی رض عَيره قلس له حرم عنڌ بی عَیلقَة ولیہ إا أن ْم نة على ذلك 


ر اة و د صدے رو در صدر وص 3 ےہ سے ؿا ورڈ ی 
ETF‏ مسناة النهر مشي له وی ليها ت ول اة َء لی أن حفر هرا فى اض 


و کے لج پھ 7۲ 


َوَاتٍ ادن الامام سوق الْکَرِیْم عندة وَعِنتمَما جف لن النهر لا تفع به إلا بالْکَریٔم لِحَاجَتہ 


کا 


لى لقعي يقليل لا ول كن فى ى دة فی طن اتر وَالی لاء الین ولیه الَقُل لی مَگان 
بعید ال بکرج َيون لَه الیم عي o‏ لير عَرَفَاءُ بالأئر 


و 4 


...ے٠‏ 
عتبارا 
ا و 
إلى الْحَریم فيه قَوقَها إل فى النهرء 
فی الیل بالاسْيقَایء وَل 


لقاع بِالْمَاء فی التهر مُمْكن يدون الْکرِیھ. وَلَايمكِنْ 


3 
لن 
س۶ ار 
َء إل بالْکرِیٔم عدر الإلْحَاقء وَوَجه اتا أن باسِْخقاق اریم تبت 


(EES ARLE DIES و پالم برع‎ 


اليد عَليه اغتبارا تبعا للنهرء ء اَل صاب اد يعدم اميحقاقم نعم کسی مت 


سے مر و 


اض على مان کرۂ اِنْ َء الله الى . 


تن : نے رش کی دوسر ےکی زین میں شب ہو امام الوعطیفہ لھڈ کے یہاں اس ےکم یں لگا الا کیہ دہ 
اس پر بیزہقائ مكکردرے محفرات صا یی ٹف فر مات ہیں اسے ض رکی ٹوک ل گیا جس پر دہ ےگا اوراس پ تہ کی کی ڈا لگا کہا 
گی اکہ یدای جات ب ےک ہہیا نے ایا ما جازنت سے اش موات میں ہرود امم وھ کے یہاں وہ میم 
یں ہوگا اورخرات صا ین چا کے بیہاں مر اشن ہوگا یوک شی رے جریم کے تھے ی ع اٹھایا جانا ہے اس ل مہ نی 
پائ کے یی اسے عل کی ضرورت ے اور عاو نے اتہر اننس او دنن ڈال کاب یماج ج اورم کے 
یر دو رین تق لک نہیں ہے لے "007 رت ہو ئۓ اس کے ےم ری ہوگا۔ 

امام ابوینہ ا کی ول ہے ےک تا ی ومارک ہے جی ماک عم جیا نکر کے ہیں او رکنم می تم نے اش 
کے ذر بج اسے پاتا سے او رکو یس می سم مکی عاج ت نہ یس م کے ظط بس میم کے لخر پان سے 
اتا ن سک کو یں میں پان یکین نخ راتفا کن ٹیس ے اور کم کے لخر پا یکین فک ںآ ہے اس لے تہ رکوک یں کے 
سماتجھ لات نکر نا مشئل ے۔ 

اور یناءی وکل ىہ ےکر ریم کے اتخقاقی سے اس پر ت ثابت موک نہ کی عمیت اتپا رر سے ہوئے اور زوا ےیک 
تول مت رونا ہے اورم کے مرم اختقاق سے اط معد وم جو جانا ے اور ظا رال صاحب اکا شاہر ے ا نیل ےمان 
ےم ان شاء اللہ یا نک ی گے۔ 
اللغاث: 

ا مسا کار کی دونوں چٹ یاں۔ تسبیل 4 بباا۔ طمضی 4 چلنا۔ ط(بطن )4 پیٹ پاٹہ اتدرولیٰ تص- 

ظاطین )4“ 1 7 ا کا ا 3ھ ۱ 
ند اور رک ر مھ 

وریت ست یی سپ کاک دوسرےکیز مین میں کی کی نرو مم وی کے یہاں ج پک صاح ب ہراس ز کن 
کی کیت پہ ہیدہ قا کرد تا اس وق کک اس ےکم یں سے ےک ج بک حراس صا ین یوو فرماتے ہی ںکہ پرا رکم تو اس 
کے لیس ہوگا کن انم نہ ری بی ضردر گی ت کرد ہاس پرچل کے او رض ہرک یحعدائی ویر ھکر سے وقت ا سکیس اس بے ڈال 
2 جس ےج شر سے 
نہرکھودیی تو امام انم ھی کے یہاں اسے ری ہیں نل ےگا ا چان ئےااء کی اماز ت سے خہرکھودکی ہو اور صا ئن چا کے 
یہاں رال میس اے مم نل گا واو اس کے یس اما مکی اجازت شای جو یات ہدء لہا ماما ام کے بیہاں جس ط رع اس مہ کل 
بش ری میں لگا ای طرح صبورت ستل یں کی ان کے ہاں رب میس موک اور رات صا یں میا کے ییہاں جنس طرح 


7 ناب جیلر(۴) GEA XR IOR‏ رز ینو ںکی کار 
یہاں ما رکو کم لگا اک طرج ورت ستل شی بھی اے ریم لگا ء رات صا کن ٹلا کی دک ےس ےکم ریم کے اخ خر 
ے فا کد و اٹ نامک ن یں ہ ےکیوکمہ پان بہانے کے لیے صا حب نملو چک کی رورت یآ ےکی اونب ر کے اندر چان ضکل ے اور 
برش رکو وکر وال ےکی کی ضرورت جآ ےکی اورظاہر ےک دور یکن یس حرج اورمشقت سے اس ےم سطرب ضرورت 
کے یی نظ رکنومں کے ل میم خابہ کیا کیا سے اک رح شہر کے ل کی کم ابم کیا جات گا اور کم کے لخ رای سے اتا 
مک نہیں ہیگا_ 

ولہ ان القیاس الخ حشرت امام م ول کی وکل ىہ ےکمراس سے پیل کی ہے با تآ گی ہ ےک تیا مو تی جرب کا 
انکارکرتا کوک ماف رکال صرف مو ر ہوا ہے نہک ہتر یح می لہا رو قیاس عا رکوتر نی مزا پا ہے کر حد یٹ 
”من حفر برا فلہ أربعون ذراعا“ کے یش نظ رخلاف تیا ی ہم نے ہی رکے لیے جریم اب تکیا ے اذا اسے غہ ر کے لے شا بت 
نی سکیا جا ۓےگا یوگ ضابط ہے ےکہ عاثبت علی خلاف القیاس فغیرہ لایقاس علیہ ن جو چ فلاف تیا ی ثابت مون 
ہے اس دو ری چ کو فیا سی سکیا جا کا ے۔_ 

ا ا فی ہووت لوا سر ےک س2 
ےرک پان ے اتفاعمکن ہے او رکنو یں می پانی ین نی راتفا کن کال ہے اور کم کے بغیر ال یوک ںیا ہا سنا کیہ 
کن وی سے پالی فیا لے کے غو ی بہت چک درکار ہے خواہ اسان پان نکا نے با بل اوراونف 7ے "ء00 
ھوانے سے راد بی رٹل فرق ےہایک کےا دوسر ےکو لاتق نیا سکیا جات ۓگا۔ 

ووجه البناء الخ ا یکا ماگل ہے سب ہک یم تل ]یل کل دی سے اس مکل یس حط رارت صا کن ےلت کی دی بی ےکہ 
جب ای موات ٹیل اما مکی اجا زت سے ہرود نے پم ثابت ہوتا سےا جن طرح صاحب طبض رب رقاب ہوتا سے ای طرئخ 
نہر کے واسٹلہ سے جریم پ بھی ا کا قبصدہ رتا ہے ادر ضابطہ ہے سب ےک جن کا تع موتا ہے اک کی با بھی مع ر موف سے اس لیے 
صا حب ضر کی بات کی مت رہوگی اود ات ہرک پٹ ل ےگیا۔ 

وبعدم استحقاقہ الخ براہام صاح بکی دل سک س کا اکل یہ کار صاح ب طب رم م کا شی نویس موک تو اس پر 
ا یکا تبص کی یل موک اور جب ت ریم را کا نئال ہوگا او صا حب ار سی ز من وا ےک تعض ہوک ادا ہرعال اس ےکن میں 
ای با تک شہارت د ےگ کہ ہے ز ن صاحب اشک سے ہک صاحپ نہرکی اور ضابط ہے س ےکہ من ساعده الظاهر فالقول 
قولہ ن تابر مال یں کے لے معاون اورشابر موا یکا قول حجر ہوم ہے او رور ر ستل مل چوک ظا ر جال صا حب ارش کے کن 
یں شار ے اس کےا یکا قول مت رہہوگا۔ 


کو رر وور ٤ا‏ برو 


و مر و تو ری سے وپ پت املك ۱ 


صَاحب رض قَضهء وله اه اَشْمه بالأُرْضِ صورتا وَتَعْی اما صورتارلاسیرائھما وَمَعی مِنْ عَيُْ 


ص وس ص 50000 


بر طر 2ھ ہے ہو ۱ے ہے 5 ؤ2 2 ہے 
یی الرس والرراعة اھر شاه لِمَن فی فی یدو ماهو اشبه به کاثنینِ تناعا فی مصراع باب لیس 


ROE STS AGS SS Ex ہے‎ 72 


فی يدها وَاليضْرَاغٌ الذَخر ممل على باب اهما يفضي لی في يم ماهو ابه بالمتتازع فيه 
وَالقَصَاءَ في م ضع لاف قضَاءَ تَرَك . 
تڑچه: اراک ہہس بترا ہوق حطرات صا کین پا کی وکل ےکم صاحب ض رکےتیضے یس ہے+اس ل ےکا 
کم ےریہ پا کوروک درکھا ای لیے صاحب ار اس و ڑن کک یں ے خضرت امام ام ھی کی ول ہے 
ےکم مم ضصورت او ری دونوں اغٹپارے ز من کے مشاہ سے دہ صصورت کے اظتبار ےلو ان رولوں کے رامک بے 
اورمتنا مشا بہت ال لے س ےک رب خرس اور زرا ع تکی صلاحت رکتا ہے اور اہ مال انیس کے ے شاہر سے جس کے بضے مس 
وچ و ”7مم کے متا ہو کے دنس دروازے کے ا ےکواڑ کے پارے میں ناکم می کہ جوان کے کے بی تہ ہواور دوس راکواڑ 
ان ٹش سے ایک کے دروازے پ لگا ہوقو ال تن کے لیے نیع کیا جا ےگ جس کے ت مس دہ چ موک جتنا زز یز کے 
زیا دہ مشاب موک اور مع اتتلاف می جوقضاء ےوہ قضا ے ترک ے۔ 
طاستمساک پچ ردکنا۔ إنقض ۲274 غر س ) راء درخت گانا۔ طزراعةبکاش تکاری- ظمصراع 4 
درواز ےکا ایک پچف۔ ۱ 
بور پالا من ےکی دوس ری ر : 
فرماتے ہی ںکہ مال میس بیا نکردہ امام صاحب اورجعقرات صا جن کے اختا فکواگ کسی کے ہیی نہ مائیں بک اسے 
ایتا اور تیا ستل مانیں تو اس ورت میں حعفرات صا یں پا کی دل ہے ہو کہ صاحب خج رض رکی پٹرکی کے د بغ رک نی 
رو کے ہو ہاور بی کے ڈ لہ پا فی وکنا ای پرقا بش مہو کی وکل ہے ای لیے صاحب ارش اس پر یک کاٹ کا سے 
اورت تی وژ ے اور لقي رشک دمل ےاورقہص ی تک س ہےء یلا صاحب مراک یکا با کک ہگا۔ 
وله الخ حضرت امام م وی کی وکل ہے ےکہمرکودہ کے اور کم صصورت اورک دونوں اتتپار ےز کن کے زیادہ مشاہ 
ےب مورت کے انقبار سے کو اس طر حک ہی ز بین جموارہوٹی ے اور ای ٹیل او بی نیس ہوتا ای ط رح ضرم بھی جمواراور براہر 
ہوا سے اورمعأ اس رع مشا ہت ےک کے زان یس جب پود ے لگا اور اک کے جاتے ہیں ای ط رع جریم اور یی مم بھی ان 
رو ںکواگانے ادر پیر اک ےکی صلاحیت ہے اذا ان حوالوں سے یم زین کے مشاہ ے اور زین بر صاحب ارک غ ے 
پا تر یی کی ای کا زی ہضور ہوک او ربچ راہ رعال صا حب ارٹش کے لیے شاب کی سے اس لیج یکا فیص لی اس کے یس ہکا 
نک صاب نہر کن می کدوک ہنم یبھی طرع رکم کے مشا ٹیس ہے۔ 
صاحب ہزاہا ں/ٹال 0 و ہو ےفرماتے ہہ ںنک ایک درواز و کے دو پٹ اوردوواڑ ہول اوران 7۰ 
OS‏ کیٹ بے ا ہواوردوسرے پیٹ کے تق وو اور دوسا ری لر ے ہوں و اس لے می اش 
ےکن میں فیصلہ ہوگا جن سکی چوکنٹ می اس می سکا ایک پٹ لگا ہوگا ال سل ہک طا جر مال ای کے لیے شاپ ہے اس لے ای ےکن 


و ناد جلرزع) تیر وہ ےی یب جم رزمینو ںک یآبادکاری ک اجام 4 
بش فیصلہکیاجاۓگا۔ 

والقضاء الخ فرباتے ہی ںکہ یہا ں تلف فی اورقا زر ہکس میس جو فیس اور قضاء سنا یا گیا سے دہ قضاۓ ترک ے اور 
ا کیل بی ےک قضاءکی و یں میں :(ا) قضاے ترک )٣(‏ قضاے کک وا خناقی _ 

0 نی ری وک ورد ن ر ر تفا ےتک می اس نمش رد 
وبرل ہوک سے اور دوسر ےکا بی تو لکرلیا چا ع ےک اکر ب قضاء قضاۓ ملک واشختقاقی ہو( جک دوصرا نام الزا مکی ے ) تو 
راس میں تھ ردوپرل ہوسکتا ہے اورت تی اس یس ووسر ےکا بی ہو کیا ہا کا سے اورصورت مل بس جب ےقضا قضاۓ ترک 
ہے اکر صاح ب ضر پٹ یکا اپٹی کیت ہونے پر ینہ کرد ےل ا کا بیزقو لک لیا ہا ےگا اور اکر وہ پد ٹن کر کنا و امام 
صاحب کے ھال صاحب ارشش کے لیے فیصلہہوگا او رخ را صا یں ےتا کے ہاں صاح ب نہ کےجقن یس فیصلہہوگا- 


رازاع فما به إمْعَمْسَاك الْمَاءِء إِنمَا راع فما وَرَأه مما يَصَلَح عرس على أَنَه إِنْ گان مستمُسگا به 
َء تهره قالخَر داقع یه الْمَاءَ عَنْ اَرٍہء الماع من ُه تعلَقْ عَق صَاجب التهُر كه َالْعَابط 


۶۶ سر ےر ھ5 و د2 ےہ ر 


لر وَلآخر عليه جذوع لاب 
زچه: اورا قدا سکوئی زا نیس سے کی دج سے پا گی رکاوٹ ہے زا5ح تو ای کے علادہ ٹس ہے جو پودالگانے 
کی صلاحیت کت سے علادہ از یں اگ صا حب ن رکم کے ف رل ایی نہ رکا پا روک د ہا چاو دوس ٦‏ وی ابی ز ن سے پاٹ یکو ہٹار ا 
ہے اورا مم مکونوڑ نے ے صا ح بتر ےج موک و( ےتہک ا یکی لیت ہے بے ای کآ دی یکی دلړار ووراک پ دکرے 
کیک ی مونو ما تک لارا ےڈ کا ما نکیل ہے اکر چ وہ ا یکی لک ے۔ 

ترا ع4 ا استمساك )را [غرس 4 اکا -ف[حائط )ديار جذ و ع4 تر [نقض پ4 ڑنا۔ 
صا ئن کی دمل کا جواب: 

پر رتقیقت ترات صا کین چا کی دلی ل کا جواب ہے جن کا ھکل ہے ےم صا ما ےلت کا ےکنا کہ صاحب پر7 مم 
اد پک کے ذ ر بی انی ہرک پان ردکما ہے اس جوانے سے ارم پر ال یکا تہ برقرار ہے اور سک قضہ ہوتا ہے ا کی کی کی 
ہو ےہ ای لیہس سپ کک اراد رسا ہے اڑا کے اس حص میس جس سے پل تا سج ینان 
اک کےعلاوہ اس حصہ یل ہے جو رکا رک اور پودالگانے کے قائل ہے اور ای کے پرصاحب نرکا یں سے اس لیے دو خم ای 
کی ایت میس داخ لنیں ہوگاء اور گر ہم تی مکی کر ں کے پور ےکم اود پو رک پٹ مز ار ےل را یکا جواب ہے س کہ 
ہا ںکھیٹیا ی ے سن ار ایک طرف صاحب نہ رای کے ڈرال اپا ای روک ر ےلو دوسرکی طرف صاحب ارش ایی ز م٠ن‏ 
شں پائی نے سے دوک د ہا ے اوردونوں کے وولوں اس پر اپٹا ن حا ر ے ہیں اس لیے اس سورت س کی ی کی کیت ای ر 


ن من قضه و إِنْ گان مله . 


7 اکا برزم) ےھ تاب لے ےو یکر 9۷00( 
ایت 0,2۶ 

ار احا کے لیے ال پ ادن یراک دج ےیل ہ ےکدہ پا صاحب طبر لاو تک ہے 
بک راس پٹ سے صاح ب نہ رکا ہن مین اس کے پ نی کا رکا تاق ہے اورنس چ 21ص/ 
ہے لک شال ال سے کے ایک کیا داز پر رتاو کک لای ہو دو دا کر زور کی کرت سےا کڑق 
رز لا کے ا یر ا کن و مت ےت ےا سے 
ا فا ےرک ی ر ا ی انت کے ںی ےا لے 
د لک نی ہوگا اور یکا فیص یھی اکس کے کیا جات ۓگا۔ 


د یھں۔ ارز ر 


لی لایع لیئر تهر یکر لی جنب مم لتر لت لتكو ارس تازه رحب مسين 
د اخدها هی صاب اض عند أب َیفیَة وا رقا هى صاب الهر خَرِیْکا مى یی 
وَعَْر ذلك وول م مکو ولیت رھ تی اھ ہو رلاطین مُلقَی 
فینگف بهذا اللفظِ مضع م الخلا . 


767627 کا ي سر ا 
زچه: بائ میس ہ ےک کید یکی خہر ہے اورال کے برابرش بن ہے اور بند کے ےکآ یکی ین ہے جوا بتر 
سے مل ہے اور تدان مم س ےکی کے لے مرا ہے نز امام ابی وا کے 0 
صان تفر مات ہیں وہ بن دنہ روا ن ےکی گی ای ےڈاس اور رکام کے سی ورم وک اور اکر وٹ کے قول 
ولیست المسناۃ فی یدأاحدھما کا مطلب ہے کہا پان شس ےکس یکا پودااورنگی ہوئ یم ی نہ داور ای اتتا سے مو 
اخلاف وا ہورپاے۔ 
اللات ٠.‏ 
مسلوی کک رھ سل وف )دلگ ی 2 لغری 

درشت ا _ 
شہرکے بن دادر پا یکی عکیت: 

مورت لے ہے سے کہ ایک ےت بن سے یراک بتر کے چچ رو سر ےآ ویک زک ے 
کل ار وع می ظا سز کے اورت تی صاحب ارش کے نو اس سورت مل امام اض ول 
کے بال دہ یت صاب اش لک ہوگی اورتظزات صا تین یا کے یہاں صاض بط رکی ہوگی اور وہ اسےٹٹی ڑا کے اور چ کے ۱ 
لیے بورکم استعا لک ےگاء اب ہنایہ ٹےککھا کاک پار تکو ہا جن یکر نے سے صاحبِ پرا یکا لص ہہ ہ ےک امام 
صاحب اورجخرات ص اشن کا رکورہ اختاف اس سورت میں سے جب ا پوس یکا ند اورکی کی کی تک کو علامت ت موی 


و ٠‏ 
و أ بھ ھچ QETE AERA‏ 
لیے صاحب بدا یآ ےک لر ولیست المسناة الخ قير لیس باحدھما عليہ غرس ونر ےکر سے ہل اور ےوضاحف 
فرمارے ہی ںکراگ رم ریم اور رصاح ب نر ا صاحب ایل ئل ےک یکافیضہہوگایاان ٹس ےکک یکا وداہوگا د پک رورت 
اختلاف سے تار ہہوگی اور کا قہ با پوداہوگا ا یک رکم کی ہوک جیا کرای عبارت میس ا یکا ین ے۔ 
کے ہے ے گ۔ ر ر9 رص ے۔ ول0 کد ر لے صھ ے ےر سو بوق روو ے5 
اما اذا كان لاخدهما عليه ذلك فصاجب الشغل اولیء لانه صاجب يَلٍء ولو کان عليه غرس لایدری من 
حر رج لا 9 ص ےرا یو“ ررر 3 2 س رس 2و ۴ 0 2 9 
عرس هر من مَوَاضع الْعللافِ أيْضاء وَکمرَة الإخَلافِ أن واي قرس لِصَاجب الّرْضِ عند وَعِنلَمُمَا 
لصاحب النهرء وَامَا الْقَاءُ الطين فَقَد قل ال عَلّى الخلَافِ: وَقِبْل ان لصاحب النهر ذلك مَالم یفخشء 
ري ووو و و دے وو ر ہو کر ےلو ت وو ٹوو ے۔ د وو کورے وہ اف 2-2 
راما المرور فَقَد قل يمُتع صاجب النهر عِندَهء وفيل لایمنع للضرورة, قال الفقيه ابو جعفر مايه اخذ 
مور کے و م ر و سارو کے ہ٤‏ د وول اھ کچ ہے دے کر نے سج و 
بقولہ فى الغرس وبقولهما فی اِلقاءٍ الطينٍ» ٹم عن أبى سف ولا أل حَرِيْمَة مقار صف بَطنِ النھُرِ 
دس TG‏ اہ رر تی 2.0 3 ہے ا ٤وب‏ ت 
من کل جانب» عن محم مايه مقار طن التهر من کل جَانب» وَهٰذا أرق بالناس. 
رچه: بہرعای جب ان شل سے کی ای ککا حر نی وغیرہ موتو شل والا ا یکا زیا دہ حق دار ہوک کون دہ یہ والا ےء اور 
ارم پر پواد ہکن ہے نہمعلوم وکس نے اے لگایا سے فو کی مواشع اختلاف می سے ہے اذش ر؟ اتطلاف ہے کہ امام 
صاحب کے ییہال ہوا لان ےکی ولا یت صا حب ا لکوہوگی اوزخرات صا ین تنا کے یہاں صاحب ت کو موی ر اتی ڈالنا نو 
ایک تول ہے ےک کی تف فی ےاوددوسراقول می ےک اکر دہ بہت زیا دہ نہ موا صاح ب غر کوش ڑا کان ے ‏ رپا مل 

رر کا نے ایک قول ہے ےکم صاضب شی رکومردر سے روکا ہا ےگا مان دوس را تو >7 ً2۰ 

گر کا نو ایک قول ہے س ےک صاح ب ن کو وکا جا گا اٹول ہے س ےکا ےکی روکا جات گا ای لی کے 
اسے ا ںکیضرورت ے۔ 

تی ابو تفر وو رہ کے ہیں میں خی کےسالے می امام م لی سے تو کو اتتا کرت ہوں اورمٹی وا لن سے تحلق 
رات صا ین کے قول لکرتا ہوں ء چم رامام ابو لوست وی سے مر وک س ک نہ رکا رکم رکے اثر فی جح کی صف مق داز سے 
ماب سے اور امامت وٹ سے مر وی کہ ہرجاب ےر کے پرےاندوری ےک مقار ہے اور بہلوگوں کے لے باععث 


راجت ے۔ 
ہے۴ 


2 
ت 


طشغل مرو نیت ید پچ ت غر سه )ا سک بویا ے۔ مر ور 4ار رنا۔ فا رفق چ زیادہ فا ےدالا۔ 


۰ 
سس 


صورت متلہ ہے س ےک راک کم بصا حب ارس یا صاح ب مر یی ای یکا نض مو یا ا علا مت شلا پٹ لدا مونو ای 
صورت میں جن سکا خرس وظیبرہ ہوگا و مرگ مبھی ایکا ہوگا کوک یڑ پودا لگا نا اود دوسر ےکا امو د ہنا اس با ت کی وکل ےک وہ 


7 ہے چلر۵) اک لاب EOE SOS‏ ریو J‏ 61( 
زین ڑپ واا دا ےکی ہی ہے ای یکل مہ ہ ےک ہم ریم پر درشت ونروت ہوں کان بی دمعلوم رک کی نے لگایا ےلو سورت 
بھی قف یہ سے مین امام انم واو کے ال یس فمرر راس SN‏ یال 
صاحبضہرکی موی اورش ر٤‏ اختلاف ہوگاکرامام صا حب مٹیا کے یہاں ال می صاحب ای ت یوور خت یرہ لان ےکا اخقیار 
ہوگا اورتخخرات صا نین بیو کے بیہاں میتی صرف ادر سرف ماح ی ت رکو ہوگا- ۱ 

وأما إلقاء الطین الخ رپا یم تل کا ج صاح ب رگوش ڈا ےکا ہن ہوک ایس تو اس سے میس دوقول ہیں۔ 
.ملک للف ف ہے چنا مج امام صاحب وٹ کے یہاں ص احب خ رور کم کی ڑا ےکا ن یں ہوگا اور صا ین 
کے بیہاں ہوگا۔ 

دو راقو ل ہے س ےک ای بت زیادہ تہ موتو رہام صا ہب اور صا ن کے بیہاں صاح بم کوش ڈا ےکا ن وکا 

وما المرور الخ ا کا حائلل ہہ س کک ر کے او رگنذرنے کے تع کی ددقول ہیں۔ 

پیل قول کے مطابقی مرو س بھی اختلاف ہے چنا چام م وی کے بیہاں صاحب نرگر ےک نیس موک اور 


رات صا یں ہیا کے یہاں ہوگا- 
روسر اقول ہے س ےک امام صا حب جلٹھط اور صا کین دوفو فر ا کے بیہاں صا حب نھ رکوک ر ےکا ےکا ای لے کا سے 
الجر کی رورت ے۔ 


فت ابو رر مات ہہ ںکہدرخت کے کے تاق میں نے امام صا حب واو کے تو لکواختیا رکیا اور یق صرف صاحب 
اخ لکودیا ےکی نکی ٹوا لے کے تلق میں حرا این ےتا کا ہم خیال ہوں اور صا حب غ موا یکی اجازت عرجم تکرتا 
7 ۱ ۱ 

ٹم عن ابی یوسف وی فرماتے ہی ںکامام ابو رسف لی کے بیہاں ت رم مکی مق داد پر جاب سے نہ کے اندروٹی ج ےکی 
منقدا رکا نف حص ہوگی سی اگ رض رکا نروف حص دس ڈٹ ہو حری مکی دار پا نٹ ہوگی ءج بک امام مھ وای کانظریہ ےک 
ج کی مقدار طرف ےم رکے انور فی ےک وی مقدار موی صا حب ہدابیفرماتے ہی ںکہامام مھ وھ کا قول اورا کا بیان 
کرد ونب روالو ںکوراحت اور ای فراہ مکرر ا ے۔ فقط و الله اعلم وعلمه أتم 


44 4 


(EET urt BEER XSF اللہ ۵2 مھ‎ 0) 


€ 
یں انل شرب کے بیان میس ہیں 


۰ 
سی 
اك 


صاحب بنایے ےکا ےک یفلیس شر ہراب ال ہتدی میس بور ہیں نہ پا مح مغر اور دی ی قق القددری نظ 
الالام خو اہر زادہ وو کاب الشر بکی ایی شرت یس آھیں بیا نکیا ےء اور احیاءموات کے بع رسای شر بک بیان ے٠‏ 
کوت ایا موات یس شر بک سب سے زیادوضردرت لآ سے اور برا نتصلوں یی بھی فصل فی المیا ہھکومقر مکیا گیا 
ہے اس لے لہ ن تصورہوح ےاور پان کی رورت زیادہ می ہے۔(عایاا/۵۳٣)‏ 

وا ر ےک شر ببس این ک لفو ی می ے النصیب من الماء ای کا حص اورشرب کے اصطلا ی ن ں نوبة 
الانتفا ع بالماء سقیا للمزارع والدواب یی کیتو ںکو نے اور جاندرو ںکہ پان پلانے کے لیے بای باری پا سی کا نام 
امطلاح شر می شرب ہے ادزشرب ام اشین کمن ہے چا 


وط مو کد ری وو ےے 9 بیو ے ور د ۶5 م تار 
ودا گان رج دوہی ار بمتع شیک مِنَ الشَفةء وَالشْفَة الشرب لی 57م وَاليَهائم. 


زچه: اوراگ سی کے پا نہ رہو اکواں ا کار ےڈ ہوق ا ںکوغخفہ سے کر ےکا یں سے اورشقہ الول اور چو پالو ںکا 
چاج 
اللغأث: 
ظبیر قاق کا ربز شفة )پا امہ چا :ید 
اش رب کا مم 
رت ار یک عکیت می ںکوئی نہر ہو یاکنواں جو یا ات او رکار یز ہو اودلوگو ںکو اس سے پان ےکا 

ضرورت ہوٹو ما لی ککو چا سے ےک وو شا الالو ںک ال سے سے رو کے اود تی حوالول لود چ یلیکو انل ےکلہ سے کے ال 
سے روکنابای تک کام سچادد انا نک راغلی تس 


٦ 


إعلمْ أن لماه انوا ع مِنْهَا َاءٗ البحَارِء ولل وا جل من الاس فبا حَقٌ الف وَسَفی الَرَاضِیٰ تی أن مَنْ 


رد ان ری تهر بنا إلى اض لم بتع مِنْ ذلك وَالإنيقاع بماءِ انحر اقا ع بالشَمُسِ وَالْقََرٍ 


راء لامع من انيا ع به على اي وجو شَاءَ ا 
ترچه: تم ان لوکہ پا کی یں ہیں ہد یکا پا ادراس مس تام لواو ںکو پیے اور یتو ں وچک ن ہے ییہا ‏ ت کہ 
کروی شس ددیاسے ایی ٹن یش ورتا چا ہے تو اسے ال سے روک نیل جا ےگا اور وریا کے اسر کرو ےا لآرا رخ 
نداد سے اتد سک ک ےک رح چا ال پان ے اتد اسل کر سے ےکوی رکا ےگا خوا ود کی 
را چاہے۔ 


۳ھ نبا بجوم و رب ڈور rei BERI‏ کی اکا ری کےا ضا چا ۱ 


اللغاث: 


مرج ماء لف ن ۔ یکر ی چ ھورے۔ 


مورت ستل ہہ ہے ب سے با سے من دروں اوردد با ں کا إل سد بہار ہوتا ہے اور جرانسالن کے لے اس پا سے ہرط رع کا 
نٹ اٹھانا اتک ہے خواہ پٹے کے فد ایل اٹھایا جاۓ یا کیت اود ہا کوسیرا بکرنے کے قر لیے استتنار کیا جائے یا اس سمت رر اور 
راس او رورا کو وکر اس ےکی می نے ما ری کی انیا نکواس پال سے استظادءکرنے سے ع سکیا 
جاۓگا ور چول رع چاہے ال سے امتا ہکرکتا ہے یکلہ بڑے ددیاک پان - عام می داق ہے اور یں طرح 
چا ند سورج اور ہوا یٹنیس ہیں اورا نکا نیٹ ہر ہرجاندارکوعام ےراہ وہ انان ہو با مدان ای ط رح در ائؤں کے نی کاش 
ھی ض بو عام اورم ہوگا اور ای کے نے ی اتا ل کر نے ےکوی بنداوررو ک یش ہو 


7 مَاء الذردية الْعظام کجیحونَ وَسَیخونَ وَدِجِلَة و وار ات» لتاس و فيه حى الِمنَة ة على الإطلاق 
وَحَقّ سي الرَاضي انَأ احبلی واحد د ارضا مِيْتَة ر ری مِنه هرا ليميا ان كَانَ اضر بالْعَامَة وَلَایَکُونَ 
اهر فی مل حو َه ماح ھی صل د هر المَاء عير ران گان يضر عة قلیْسَ له ذلك. ي 
دع اضر عنقم واب ذلك ين أن ل إلى هذ لجاب إِذا الْكسَرت ضِفتة فْغرَق الْقررى 


ےج ہج ت 


ورای وَعَلی هدا صب الرّخی عَليْهِلَنَ سی التهر خی گخقه لاسي به. 
ترچه: اور دوسرئ یمم بی بی دادیوںک پا ہے جییشکون تو ند جل اورفرا ت کاپان چائ یں کے لیے ان مس پینے کا 
کن ت ی الاطلاقی ے اور زینو ں کی سین ی کا ن اس طور ہے موک اک کروی قش اض موا کا احا E‏ یی ابت 
ٹہ کھورے نو اکر اکا رہل عوا م الناس کے لمرد e‏ 1 کیت ن مو( تو ی اراصی کا کی کن موا )اس لی کہ ہے 
وادیاں میا الال میں یل 97 س0) اکر یسک یل ۶ا م کے تسان د ہوا سے ر 
کنودن ےکا نیس ہوگا وم نزو کا واجب ے او رر راک صورت مل نے 0 ال طرف ہہ پڑے اکر واو یکا 
کناروٹوٹ جاۓ اور بستیوں اور زمیتو ںکوخر کر ڈانےء اور اس عم پر اس بیس پین کی لگانا ے یدنہ بین کی کے لیے شب کنا 
نی ی کے نے اس ےکا ےکی طرح ہے۔ 
اللغاث: 

لادی وادیاں مراد دیل ل ۔ وإ ضقہ کنر وڑقر یئ متیاں۔ ور حی € کی شق 64ن پاڑن۔ 


9 آنا ہل جرد سس SERE‏ تر زینو ںکیآادکا رک ام ۳ج 
پک دوریم : 


صورت ستل ہے ےکہ پان کی ووسر یتم بئی ڈگ وادیوں اورضبرو ںکا پان ہے کے نپ کون کو نوجل اورفرا تک پان 
ہے اس ی نی کے تل لوکوں مو کیل ہی ہکرس ہش سے ہر کے لے پاد ہکان سے٢‏ پا تر ای 
سے زیو ںوی اوراس سے تیرو غیرد کا لے کات ا کا کم می ےک ہاگ راس تہ ر سے بای کا لے او رض رکھود نے می کوام الا یکوضرر 
بی اتہک یک زین ےکوی چاے ایک سورت میں تزا وادلوں سے زین سنا پائ چ اورن یش رن کوک مو 
280 سے دد یا کا کناروٹوٹ جا اورا ی پا کی بستیو کو چاو وبر پا وکر سے اس لی ےکی کے لیے ایا کر درست . 
یں ےک وا سک مت ا کو زی ہووم دور ےکی زین شی نہ مونو ایک صصورت میں 
زمینو ںکواننا بھی چا ت سے او رض رکا لٹا بھی درست ے۔ 

وعلی هذا الح فرماتے ہی ںہ اس یحم بے رکوہ وادییں سے پین گی لگا ا بھی سے سکن اکر بین کی کان لوکوں کے لیے 
نعمان دہ بوت درس ت یں ے او راگ رحتصان دو نہ ہو وکو مر یں ے۔ 


الات إا حل الْمَاءُ فى امقام فَحَقٌ الس ابتء وَالصُل فيه ي َ9 الا الناس شرگاءُ فی 
ڈلاٹء فی الْماء ء والگلا واتار را ينتظم المرب وَالشرتٹ خض مه ال وبقی الان وه الَف 
ورلن اليْرَوَنَحْوَمَا ما وضع لِلاخْرَاز وملك الما بدن لطبي إا نکش فی اَرضٍہء ون فی اق 


م 
GF‏ وو 


الشفة ضرورة ن الإنسَان لایمکتا اہ إسُصحاب إلی کل گان وهو محا إل لته وهر فلو مع 


نی لی حرج عو رر رت ا اتا کو راغي اهر ن تزا cé‏ 


د کے9 ا 


اضر بهم او لم يضر ره خی حاص لهم رلاضرورة وَلانالو أبَحتا ذلك لقعت مه فعا لشب 
تنجد: اورتیس رینم ہے ہک جب پا مڈارے میس دائل ہوجاے ےپ ےکا ن جابت سے اوراس سلسلے ی سآ کا ہے 
فان اکل ےلوگ تن چزوں میں شریک ہیں پان مھا او رآگ میش اور ہے عد یت شرب اورش رب دوفو ںکوشائل چ کن اس 
0 .۶,۷ 0+ لی ےک ہکنواں وظیرہ اراز کے لیے موضو یں ے اور 
اراز کے بقی مو یں ہوتا لے ہن اگ یکی زین می ںسگکھربنانےءاورال ل کہ پی کو با رکٹ می ضرورت کیو انان 
کے لے یک پا سات رکا فیس ہے ج بک اہ ںکواپے لیے اورا سواری کے لیے پای کی حاجت چ اپزا اگ راسے پاٹ سے 
روک دیا جائے یتر لی رکا سیب ےی راگ رس ینس نے اس پان سے اپٹی ای نکوسیرا بک ن ےکا اراو ٥کیا‏ جن کا اس 
نے اح کیا ا ہروالاں کے لیے الف کو کم سے رو ےکا ےنوہ ران کے لی نرہ یا سرد ہو ای کہ یا ن کا 
نان ہ(اورباخ کک ےک یکوئی رورت یں سے )اورا لی ےک اگ م نے اسے صاع قراردے دی و ےکی مشفعد وت 
0 


7 نا بل جلر(م) AERA DIE X‏ ریو سک اور QEL‏ 


# 


اللغات: 
کاڈ پا ر ہما ۔ فاظبی پچ رآن۔ تکس ) بعٹ بنا نے۔ پا بنا )ا لوطلا ل کروی ۔ 

9 رواہ ابن ماجہ فی سننہ 9ء 30 
تیر | 
ال عبارت می پان کی تی ری مکابیان ہے جن سک حاصل ہے ےک اگ رض راو رکنومیں ویر وکاڈ ارہ ہوجائے اور دہ پال کسی 
کے جے میں دائل ہو جا تو ہنی کسی کو پیٹ س ےکی دو کےگا الہ زی نکوسی را بکرنے سے دو کےگا ہیوک صد بث پاک یں 
ہے لوک تن چچیزوں س ش ربک ہیں :(ا) ی س (۴) نگ مس ٣(‏ )گیا ی جس اور مد یٹ پاک میں اکر لفت شر بآیا ے جو 
شرب( پا یک حص )اورشر ب ( پان پچیا) رولو ںکوعام اور شای ےکن پا انا اس مد یث مل لفط شرب سے شر بکو خمائ فک رلیا 
گیا ہاور بن پیک نہوم ا ہے اوراس سس بک شرکت ہے۔ 

ان مل ی تی رمل ىہ ےکک وی اوروادئی دغیرہئیش جو پان ہے وہ اراز کے لیس سے بک میا الال ے اورمیاح 
ال سکام ىہ ےکا کا اتال عام ہوا ہے او ری کے لی ےکوئی پاد نیس ہو تی اپا صو رت ستل شک یکنو ی ویر ہکا پا ہر 
تس کے ین کا اجازت موی ا کی مثا ل ہیں س ہک یی پر ےک یکی ز من سکھ اق جن بتک صا حب ارش ای 
ہر نکو چک ر ا کا اترا زی کر ےکا ای وقت بن ماع الاصل اور عام الاستعال ہوگا ای طرں حکنومیں وغی ہکا پا فی بھی جب تک 
صاحب یرک طرف سے رڈنٹیں موک ای وق تک مہا الاستمال ہوگان---- 

ولان الخ تی ری ودل بر ےکانان یا زنر یش ن کا بہت بو اکل ل ے اور ای کے اغیرحیاتی انس ای کی تاتا 
ےا لے انپانا نک رورت ے اور جرگ انان ہمروشت اپنے ا ای کی رک اتا اورو وسر ویره کے دورا نکی 0 
پینےکاتاع ہو٥‏ ہے ال ےک کی انا نکد پیے کے پان سے لکیا جا ےگا ور ضتر سی لازم ہدگا والحرج مدفوع فی 


فان اراد الخ ا کا عاص٥ل‏ ہی ےک ہاگ رکو یس کی کے صے سآ سے ہوتے پائ سے ائ یی ار موا تکوسیننا چا سے 
صاحب ماءاورائل شرکو یق ہوگا کہ وہ ا کوکا م سے باز رن ہکیوکہ را نکا اپات ج اور ا سے © نی کو کے 
ٹوک الج ئل ے اور 7 یہاں یکول رورت کی یں ےک وچ ے پال یکو میا کرم طروری ہو لپڑا 
بلاضرورت ا کی اچاز ت کٹل ہوگی- 

وَالرَابع الْمَاءَ الْمْحْرَر فی الاُوَانیٰ واه صَارَمَمْلُرُگا له بالاخراز وَانقَطع ق 2 ٥‏ عَنَه كُمَا فی الصَيْدِ 


6 م 94 ہیی 2 


7 : 9 اس وس ت 0- ٠‏ : 
اروا یت یہ م لرگ تعر لی الال وو ما روا علی او سرک سان فی تزیم وز 


REE RL DIL! ر آفال‎ 


ول دئعے ۲۱7ر 


جود وهو یساوی نصابا لم تقُطع يده 

رچه: ار چیم دہ نی ے صے برنتوں می ںکفو دک رلیا گیا ہو اور ارا ز کی وچ سے وہ اس کا لوک وی 2-2-7 
وسر ےکا تفع ہوکی ہو کے چ سے ہوۓ شکارم لیکن وم لکی ط ر فنظ کر تے ہے اس میں شک تکا شرموجود سے اور 
دعل وک ہے سے ہم روا تر گے ہیں > یہا ںک کک اگ ری انان ےکی ایی کہ ا کی چود کی جہاں پان کا ایا جاک ہو 
اور بای نصا ب( رق | کے برابر موتو بھی ان کا تج کی کا ٹا جات ۓگا۔ 


اللغاث: 


محر ز وکیا ہوا زنر وکیا وا۔ ا وانی م4 داعد انب من طاصید )غار یعرز عق _ 

فرماتے ہی ںکہ پانی کی چوک کم ماہجرز ےکن دہ پانی سے جے برتتوں میں ک رک رکفو دک رلیا گی ہوا کم نیہ ےک یہ فی 
کے وا ےک لوک ہوچاتا ہے اور دن رلوگوں کے میں معدوم ہوجاتا ہے می درتو ان کے لیے اس پا یکو پیا چان سے اور تی 
دوسرےکام بیس لا نا کے کار ج بت کسی کے قضے می نیس ر ہتا اس وق کک وہ مہا الاص٥ل‏ ر ہتا ےلان ج بکوگی ا سے کپکڑ لیت 
ہے نے پچھردوسرو ں کا تن اس سے سے ہوجا جا ے۔ چون مارک بیا نکردہ عد یٹ الناس شر کاء فی ڈلاٹ الخ کی طرفنظر 
ES‏ وا ض دن EEE A LE EKE IE‏ 
کر ے جہاں پانی شک لل پا ہو ا کاپ یں کان جا ےک اہ چ ہے ای نصا ب رہ ن دس درک مکی مالیت کے برام مو 
TO‏ وان میں شرت اور استختقا کہہے موججود ے اور شی ہ ہکی وج سے عدساقط ہو جا نٹ فقہ کا بہت 
بور ضا ےک الحدود تندرئ بالشبهات_ 


7 رد سپ گڑوے وصےء ےد‎ ٤ دو‎ ETE 
ولوان البير اوالعَين أوالحوض و عك جل أن بتع ن ہہ بی فى يك ا‎ 
ا گان يَجِد مَاءَ خر يرُب مِنْ هدا الْمَاءِ فی غَیْرٍ ماحد وَإِنْ گان لا جد يقال ِصَاجب التهر إا أنْ‎ 
تَعْطيَة السَفَة وتر گه بَأَخَذَه تفه برط أَنْ لا يَكُسِرَ ضِفَتةء وَهٰذًا مَرُویٌ عَن الطحاوی, وَقِیْلَ ما قله‎ 
E ظ2 ا 9 رد گھ 22 ر سس 9 رع‎ 
اذا اح ارط گول اما إِذا اح ارط موات ۱ > لا‎ 
صَحیح فما إا اتفَرَ فى اض مَل ذا احتفرهًا فی ارض مَوَاتٍ لیس له ان یمنعةء لان‎ 
نے و‎ e ٹرے ہے ےر وار ٹر رٹھ‎ 
مراك كان مشترکاء والحفر للاحيآء حى مشترك قلایقطع الشركة فى الشَفَة۔‎ 
تنجد: اوراگ ری کی کیت س ںکتواں یا چچشمہ یں یا مہوت اس بیط کہ بان ی دانےکواہتی کیت شس وق‎ 
REE a کے سے روک د سے جب پال پےے وا ےکا پالی کے قر یب ووسرایانی یر‎ 
لر | موتو ہروا سے س ےکہاجا ےگا ی تو تم ازخود ا سے پان پلادو ا ا سے چھوڑ دوو ویز ات خود پاٹی فی لگا ان شرط کے ا کے‎ ۱ 


0 1 بر EAA DIOR‏ زیو ںک یآ باوکا کیا ےےاضام چر 
دوض رکاکنار وی و ڑ ےکا اور پرامامظحا وق موی سے او رہ امیا ےک امام یو یکا با نکردوقول ال ںصورت کت ےجب 
اس نے اپ موک ہز ین می تر ویر مودک ہو 

یکن اکر ای نے ای موات می سکھودا مولو ا ےش کر ےکا فیس سے اس لی ےک موا ت شت ر کی او رکنوا سکھودنا جن 
شک کےاحیاء کے لیے ہے ا لیے لپن ےکی شرک تک فی یکر ےگا۔ 
طبیر 4 کواں ۔ جڑعین 4 شس طلاحوض )۳لا ب۔ لاضف ہکنارا۔ احفر بچدکھودنا۔ 
کل وک ز ین سک ےکٹو مس او رش رد نی رد سے شر بکا فی : 
ورت مستلہ یہ ےک ہاگ رک یٹ کی لیت می لکنواں ہو یا ضب رہد یا جو جو یا ال کا چشمہ ہواورای نے اسے الوک 
رین میں تھورا مونو اسے بین س ےکر دہ ووسرو ںکوا یکل وک ز مین می سآ نے اورا شردردے 0 ہے نے رواو ے اش لہ 
اس کے ری بک ف رلوک زین اورنپرٹس فی داب ہو بین اکر ا کی نہر ویره ےآ ی پاس پان کول دوسراذ راو تہ ہو 

اورک لکو پان ہیی ےکی ضردرت ہوقذ صا حب ٹہ رس ےکہاجا ےک اک بعال ی و مازخ دای پیاس ےک با پلاذد یا اسے ابی زین س 
آک پا ی پٹ کی اجازت دبدداور پیش رط لاد وک و وشار لکل ز قصا نک کر ےگا صاح ب پرایی فر ا سے ہی ںکہ ہیا عحاو یکا 
یا نکردوقول ہے اور اک صورت یچ ہے جب خبراورچشمہ وی یٹس نے ابی کیت می ودا ہوا جیا ک شرو رئ یس اہی کے 
مطالق م نے وضاح تکی ےکن اکر کی نے ارش موات می ںکتواں وی ہکھودا تو اس عصورت میں ووی پیاسے ا پالی کے 
ضرورت منبش لوا سے روک ےکا تزا رک ہوگا کنل موا تق مرک ےاوراں می سکنوا ںکھو رک رح مخت رک ج یکا ااءگیا 
گیا ےپ اس احیاء سے دوسرےلوگوں کے پان ین کا اتان ٹنیس ہوگاء بک ہررکی کے لے اس مس اقل بہونے اور انی نے 
801 2 


ر رہ وہ و ا وہ 7 9-2 دہ 7 ا وم کے 1 و e‏ ۳ کرای ہے ص کو 7 می 

ولو منعه عن ذلك وهو يخا على تفيه آو ظهره العَطش لَه أن اله بالسلاح» لان فَصّة إتلاقّه بِمَنع 

رظ رور اوت و رت ہج 2د رر فک بود یئ یہر 7 آ7 ضس ۴ ا سر 2:3 اتل ا 

حقه وهو الشفةء والمَاء فى البیر مباح غير مملولؤ؛ پۓخلافِ المَاءِ المحرّز فى الإناءِ یٹ يقاتله بغير 

ب 30 سب سر ۶ تس 00-0 یھو سثچر ر‫ 7 ےگ ھب 3 0-7 اسان 

السلاحءرلانة ملكه وكدًا الطْعَّام عند اصَايَة المَحمَصةء وَقِیل فی البیر وَنَحوهًا الأولى ان يقَاتلَهُ بير 
3d‏ 


ےڈ ر دص ہے ےد رت سر سے سے رح حر کو یو 
سا بعصاء لانة إِرتکب مَعصية فقام ذلك مقام التعزیر لَه . 


زچه: اور گر صاح ب شر نے پیا ےکو اف نے سے روک دیا حالا لک اے ابق ان بے یا ای وار بے پیا یک خوف ےا 
پیا ےو برت ے وہ صاحب ماء سے تیا ر کے ڈر تا ل کہ ےہ ای لی ےک صاحب ما نے اک کے کو رو کر اسے پلا کک تا 
ابا سےا را کن چیا ہےء او رکنو ری کا پا مباع کوک یں سےہ برخلاف اس پا کے جو تن میں بر لی گیا ہو چنا یو تیار 
کے فی فا کر ےک ای ےی ےک گھرنے والا ای ای کا کک سے او رتخصہ کے وف کیا ےک کی می یکم ےء اور ایک ثول ہے ےک 


3 انْالبا جلر(م) XIO‏ فیا یک نمیو ںک یآ ہا دکارکی کے اکا م 4 
کنومیں وغیبرہ میس جتھیار کے خی رای وغیرہ سےا لکرنا اتر ے: ای ل کہ صا حب طبر نے می تکا ارا بکیا ہے لپا اش 
کے نھر ےتا مقام ہو جات گا۔ 
طٰظہر ہو سواری ء جانور۔ ططاعطش 4 پیا سلا ح )یں ال ل اتلاف 4 بلا ککرنا۔ إامخمصة) نات ۔ 
نپ بن بعصا 4لانی۔ 
پیاس ےبڈ ور باز و فی لی ےکا کن : 

صو رر مستلہ ےس ک اکر صا حم ماء پیا تو پان د سے سے انیا رکد ے اور پیا ای شدت ےکی ہکم پان نہ پیٹ کا 
صورت یس انا نلوا نی یا اپٹی سوار یکی ہلا تک خرش ہولو اسے بین ےک وو موا رکا نے اور صا باء ےطرے وت 
کیہ صاحب ماء ال خطرناک پوزیشن بیس پال تہ دس ےکر ا کی جان ینا چاہتا ے لہا ای کے لخ ےکی چان مار نے جیما ہی 
متام کیا جا ےگا اور ا کا واد راست قال پا لیف والسلاح ہے گوگ ا کا بای جب برشن ویره کیل ہے او رکنوبں میس ےلو 
اہر کہ وو ماع ہے اویل کی ے اورمباح چیڑرے روگنا درس تگال ہے۔ 

اس کے برخلا ف اکم پان بن می سک ریا ہواور پا کی می تا زک سورت عال مولو بن دانے سے بھی ز وروز یرد یکر کے 
لیا جا ےکا ہم اس ےتال بالسلا کی کیا جا ےگا یوگ بن میں کر کی وجرسے بین یتین اس پان کاب کک ے؛لبذا 
ا کا جم صاحب بی ر کے جم کم ہوا ای لی اس کے سا تما می اوت ھی ےکا م چا لیا جا ۓےگا۔ 

وکذا الطعام الخ فرباتے ہی ںکہ جم پان کا ہے دج یکھانے کا بھی ہے اکرکو ی سکئی و ںا جوکا ہواورشدت بجو کی 
وہرے پاک کے الم میں بواورجش ننس کے پا ںکھانا و وہ دس کے لیے تار موتو ال ےکی جب راد رق ا کھانا لے لیا جا ےگا 
اورکھو ک کی چان چا جات ۓےگی۔ ۱ 

وقیل الخ ا کا عائصل ىہ کم نے مکی سورت می صاحبب بی ر کے کر نے پر اس سے قال بالسلاں کا م دیا ہے 
ا عم یس بتر ہے س ےک قال بالسلاج کے میا سے قال بالتصا حن لای ڈت ے سےکام چلایا جا او تھی رنہ استعا لکیا جا ٠‏ 
ا ای ت وکر وو محصی ت کا اراب را اورم تس محصی تکوزج در کے مزا دی چان ے اور لاشھی زج وق 
کے کن وائی ے۔ 


7 ادا کا“ 2 f‏ أ اس ٤ر‏ 239 اور گے ہے وو و و یہ او ہر کک ےر ا سے 5 2 کرس ر 
5 ا ۰ 1 : + : 
والشفة اذا کان ياتى على المَاءِ كله بان كان ججدولا صغيرا وفيما يرد من الاب والمَواشى كدرة ينقطع 
کو و موا 3 ۳ ارو 2و 2 و سر ےو گت کے بے 322 ۔ رر ے ڈور ہے رور رو9 لئے تھے 
الماء بشربھاء قیل لايمنع منهء لان الإبل لايردها فى کل وَقپٍ فضار كالمياومة وهو سبیل فى قسمة 


¥ ا وو 2 


سر f‏ س ھی ا EHS‏ 2 2 ع س I‏ 
الشربء وقیل لَه أن يمع اِعِبَارا پسّقي المَرَار ع والمستاجرء والجًامع تفويت حَقَه» وَلّهم أن يُاخذو 


وہ چ 


ہے ر 7وا ۰ سے < ہے کے ہے 7ھ رد ےے۔ 2 2 
َء من الوْضوءِ وَعَسلٍ الاب فى الصٌحیٔح لن الم بالوضوء وَالفْسٍِ فيه كما قبل يوذِیْ إلى احرج 


و ناب بل کل کڈ AERA‏ ریو کی ارک کے اکا ا 


EPP 


وهو مدو ع . 

رچه: اور پان بنا کر لیر سے پال کوٹ مکردے پا بیط رک وہ چھوئی کی نای ہواوراوٹ اورمو یٹ یکرت ےوہا ںآے ہوں 

ن کے پنے سے پالی ضتم ہو جائ ےت کہا گیا ہے ےکہ صا حب ماء پان بے سے کر ے »وتک بمروقت جانو رآ تے لپا ہد نکی 

اگ قر رک رن ےکی رع وکیا اود شر بک خی مکا ایی ط ریت ہےء اود دوس راقول ہے س ےک ہکھتقوں اورد رض ںکوسی را بک نے بے 

تیا کرت ہو اسےے ت کر ےکا ہے اور( تیا یکی ) عل جامعرال کےا نکینقویت ہے۔ 

اورلوگوں کے ای نکی سے وش واو رک ڑے دو Sa‏ ا 0 لین کمن ے یوت نای ہیں وضو 

کرنے او رکپڑڑے دع وکام د ینا چیہ اک کہ گیا ےی الی ارح ہے او ررر کو دو رکرد گیا ے۔ 

اللَات: 

يۆجدول )انال چون ہر ابل اٹ - میاو مة بارکیکاون متررکرنا- 
1 م ہے کے اند ہل کے مقر ہے سے حکرنا: 

مورت کل ہے ےک ہاگ صا حب ما ءکا ای کی چون نی لجع ہواوراسے مہاند یشم رک اونٹ اورمویشیوں کے پال ہے 
سےا کاپان م مو چا ےگا نواس رو کان ے پا کں؟ فرماتے ہی ںک ا یسل میں دوقول ہیں: 

)0( 7 ا سے یدلہ اوف وره ہے وٹ 7 ےَ کت نون جاے لے دن س ای فآ د مر ی 
جاتے ہیں ء یادن یش ایک مرجبہ ہے سے ا کا انی م ہیں ہوگا او ری ط ررح د نکی ارک مقر رک کے بف پلانا درست اور جم 
ہےاوراس بای می لک یکو مع مکل یں سے ای طرح صورت مسل ہی لبھی صا حب اوا کس حاصل ہوگا۔ 

(۴) دوسا قول ی س ےک رج ط رح وو اس نکی سے دوسرو ںکوکحیت اور درخ کی سیا ےک رکا ہے اور ا ےن 
مع اسل ہے ای رع دہ جافوروں اورمولیٹیو کو پان پلا نے ےگ روک سکتا ےا سے اس با کال افقتیار ےکور کے 
کیت ویر ہ یت ے ا کان یجن پان ت ہوا ای طرح مومیٹیوں کے پینے سے بھی ا کا ن تم ہوگا اس لیے مولیٹیو ںکو نی 
پلانے سے روا جات ۓگاء الہ عوام الا کو تہ پا ہے سے یا ۷٣۷۷‏ ۶ !٭!ە, ےدعو نے کے لے فی لے سے 
ردکا جا ۓگا یوگ نس طرع ہے کی عاج تن ہے ای ط رح وض وک نے او رکیز ے رکو ےکی عاج تبھ ینف سے ءا انی ے 

کر وضوکرنے او رپپڑے دھونے می سکوئی حر خ نیل ےہ ہاں نالی کے اندروضسوکر نے او یڑ سے وو ےکی نحت موی »کیو اس 
کے طخ می N‏ 
امو رک اجاز ت نیل ہوگی الہ الگ سے پان ےکر وضوا ور کل شیا بک اچازت ہوگی- 


٘ 
1 س 9 


و إن اراد أن مَسْقیٰ سجر أو ضرا فی ڈارہ حَمْلا بِجَوار؛ له ذلك فى الصَّمٌء لان الناس يَوَسَعونَ فيه 


ويعدون الع مِنَ الدَنائةء ولس لَه أن يَسقى أرَصَه وَتَخلَه وَسَجَرَه مِنْ تهر هلدا ١‏ الرجا 


En 
یا‎ 

O 
0 
ا‎ 


(IE LTE OER SF وٹ املع برم ہکم‎ 

ےو ری کہ ےط ا کے ور رھ رد ری ہے لے و و ٹاو و سیک و 

مس سیت پسشر سے سو سو بس یہ 
ی رہ موہ را ہگ سے نے ت ہس ود ر و 

رہ لع درب عاج ران ليجل حل اجب ار » وَالیْفَة تَعلَق بها حَقَه حه لایمک نه الیل فيه 


رش و > 


وَلَاشَق الضفًةء فان أذْنَ 1 صاحبة في ذلك رَاعَارَهُ قاباس به» ل حقة فتجري فی یہ الابَاحَة کَالْمَاءِ 
المُحُرز فی إِنَائه. 
آ۹ : اور رکوئ یٹس ا ےک رگ رک اپ درخ تکو یگ کی لوار سینا پا ے تو انس تول کے مطابق اسے بین ٠‏ 
ال ےوک لوگ اس یل فو ےکا م لیت ہیں اور ےک ےکوکیینہ غا رک کے ہیںء الہتہ اسے ال ںآ د یک خہر سے اس کے 
کو یل او رکا یز سے اا لک ص رع اجازت کے بی اپئی زشن ا مجور کے درشت اور ویر ورخ کو می کا نی ہے اور صاحب 
واا سے دوک کان ہے ؛کبوککہ جب فی ہڈارے میں وال ہہوگیا و ہریک کے لے شر بکی رک شیع ہوئی اس لک 
(اب )شر بک با رکنے میں صاحبیِظمر ب کر ب کوٹ مکنا ہےء اور اک لے یک سمل صاحب نرکا تت ہے اورضہ ر کے 
گتار سے ےکی ا کک ملق ہن ددسرے کے لیے ندا یس میں پانی بہاتئمکن ہے اود نہ یکنارےکو ہیا ناکین اکر با کک 
نے اسے ا کا مکی اجازت د یرک اور اپٹی شہراسے مسمتعارد یدبا تو اس می سکوئی مر ج یں 002 ہے لبذرا اس میس 
اا حت جار موی کے وہ پا فی ش ےکی کے بین می کرد گیا مو ۔ 
اللغاث: 

لإخضر )ہزرہ حمل 4 لادنءاٹھانا۔ طاجرار پچ داحعد جرگ ے۔ و دناء 3 مکی _ اقا کر إضفة) 
کتارہ۔ عار ق ی4ا لکوادعار ےد ےدیا۔ 
کک دوسرے کے باس گر ےھ رکے نے جانا: 

صورت مستلہ یہ سب ےک ہاگ رس یکی تا فی سے دوس اش اپ کے ا گے اکان ویره می پا جرب رک را ےگھ کے ورضتوں 
ا چاوار یکویننا جا ےت ا تول کے مطابقی اسے اس ام رکا عق ہوگاءکیوکہ پان کے جوانے سے اس طرح کےکاموں میں لوگ 
AENEAN‏ ای ےک ود د ا لک اجازت 
ہے اورضابطہ ہے ےکہ الطابت بالعرف کالغابت بالنص ن جو چ غرف ابت ہووو نصا اور سراحلا غا بت شدہ کی ط ررح ہو 
ے اورصراحتا ابت ہو ےکی سورت میں صا حب ماما مع مال یں موتا پار ثابت شد ہ ہو ےکی صورت می کی اع 
کر ےکا یں ہوگا_۔ 

ولیس لہ پال اکر وہ صاحب ر چڈ ھ ہا ہیں اور یٹ کی چک سے کے بعدسون کابھی پلان بنا شن انس فی سے یا ای کے 
لاو کی کک ےکنومیں اورا کی تہ ر کے پا سے ابی زین یا انا یت وغیر ینا ا ت ج بکک صاحب با ہک طرف ےصراح 
اجازت نہ لے ال وق تک میں رک ہوگاء او رار صاح با بء ای سے ع کر جاے ےا ےگل ایر ہرک لوا سا 


72 الب بلر) EAA DEIR‏ جر زینو ںک یآ بادکارکی کے اام 4 
نے ا کے کی ی ان یر تین اھ ری کا ات ےی ا 
سے ا مان کک وت وگ جر درست یں ے۔ 

ولامن المسیل الخ فرماتے ہی ںکہ اس لس کی دوسرکی وکل ہے ےک یل ن پان ہی ےک چ اورب پاوغیر کی صاحب 
نہر یکی لیت یس ہے ادر بل رکحیت ویر ہکی نیا کے ےہ رکا جھکنارا کا ٹا جات ۓےگا اس ےبھی ا سک تلق ہے اب اگ رہم 
ف ا اک رچھی دی نے پچ ری وومسیل اور ضعت اہر س کریش جات ےگا اور ما کک ضس رکی اجازت کے !خر 
ا کی یل سے پالی سے جان ےکا حت رارک ہوگاء ہاں ار صا حب ٹہ را سے ا کا مک جات دید ے یادوضراسے ستتعا رد یھ ےت 
راس ںوی ورل ہے اس کے کا ونر ہکرنا سب چائۂ ہوگ ای لیے وہ اکن اورا کی کیت ے اپا وہ ی 
کے ییے چا ہے اسے میا رکا ہے جیسے ار کی کے ب میس فی را ہونذ دوسرے کے لیے ا کی اچازت کے !غر اے استعال 
کرنا درس گیل ہے لان بین واک رقن س ےک وہ ی کے لیے پا سے اسے مرا ںکرسکنا ےہ اس ط ررح سورت ستل بش 
صاح بن مکی ن کروی کے ج جا ہے مبا کر دے۔ فقط واللّه اعلم وعلمه اتم 


454 4( 


او رب و AERA SDS OSS‏ ٹھج 


ان E‏ لے 


صاح کاب واو ما شرب ت بع رگ ری اا 2 یا نکر کے اشارم دےرہے ہی کی کی صاحبیشرب 
کون رکھودن ‏ ےکی رورت ںآ کی ہے اورا ہلل ٹیل ارف وره ےئ پا تناز ع وتا ہے ا لی شج رہ تہ رہ کے سات سے 
اتی ت رو رک ےت کہ بروفت فت ہوا رکا سد با ب کیا چا کے _ 


لو رتو سا دو ردو روڈ راو رو گ و 
قال رضي الله عنه الاٹھار تادئة: ٠‏ نهر غیر غير مَمْلوك > ڪڍ وَلميَذُعل ماه فی الَقَاِم بعد ارات وخوم 
مدق دار4 ہے رع او عوھے د4۶ 


ونهر مَمَلوٰك دَخَل مَاوٰهُ تحت الْقَسمَة إلا أنه ام ھا فصاو رف 


9 7ے سر ر ای 


رَالقَاصِل بيتَهُمَا إِسْمِحْقَاقٌ الشفعة به وَعَدَمه. 


تر چه: ساحب بدا بو فرہاتے ہی ںکہنبریں تی طر س کی ہیں کیل وغھ جو کس یک ینھلوک ہواور نہ تی اکا انی بھی 
تک ہڈارے مس وال ہوا ہو ہیی شب رفرات ویبرء دوسرکی دوضہرے جس یک یکملوک ہو اورا ںا انی بھی ٹڈ ارے میں وال ہوگیاہو 
روو عام بو کبری وو نہر ے جو یک ی مارک ہ+واور ا کا پای ھی بوارے میں اقل ہوگیا +واور وہ خا ہواوران دولوں کے 
درمیان عدف “ل اس کے ذر بیج شف ہکا ا قان باعدم اتتا ے۔ 
طمفاسم چه کی ۔ طفاصل )دہفر۔ 
خبروں گی اقام: 

صاحب لتاب نے ال عبارت میں ض کی میں یں بیان فر مکی ہیں (۱) یی م ای نرک ے جو نہ کس یک ی موک ہواورنہ 
بی الک پا کے اور ڈ ار سے ک ےت دافل ہو بک جو ں کا7 تول پر ان بت ےت نے گل اجازت ہے 
رات شبردجلاور ہمادے یہا یہا ںگگا )چ کک کوک باورا کاپان کی یم شد ہو تام 7 
خی توم یا جماعت کے لیے نہ ہو بک الاعلان با الاستحال ہو( ۳) تس رب یم و نہر ے جیلو بھی ہوا سک انی بھی شدہ 


8 0 
1 اہ 7+200 SF‏ بجی REE STS A‏ 
ہواورو کس لصو تو مم او صو برادریی کے ل ےننس مواور ہ کیا کے لیے اس میس منہ ار ےکی ا جات ت ہو 
والفاصل الخ فرماتے ہی کش لوک عام او رض مملوک نای کے درمیاان حد فال ہے س ےک اگ اس نہ ر کے ر یت 
: صاح ب نہ ر کے لے شف ہکا ا خاش خابت ہو9 خاصس سے ودنہ عام ے۔ 
7پ 2 ےد ر 20٤‏ دہ ر ڈو و 0 کے 3 وو بس و f‏ کو II9‏ 
قالاول كرَیَهُ على السلطان مِن بيت مال المَسَلمِينَ لان مََقَقَة الگری لهم فتکون مونتة عَلیهم وَیصرف 
و 3 7 2ے پ2 و و لو 6او و 26 ت کا سے تھے پر 0ج2 ر + ود ید ہڑھ< 
اليه من مُوتجه الحَرَا ج وَالجزيّة دون العسوْرِ وَالصّدقَاتِء لن الثاني لِلفقرَاءِ وَالاوّل للنرًائب» فان لم يكن 
رہ 27 اف پر 3ر رو و سا ا سا پت وک ا ا وو 9ر 0 2 : 
في بيت امال سىء امام جير الاس على گريه إِحْيَاءٗلِمَصلِحَة العامة إذْهُم لاقيو نها بانفیِهِم وَفِي 


ت 


و واوو ای و 3ے ر ر 


۱ 
مله فان عُمَر ل لت رکم لم رلاد کم اه حرج له من گان طبه وجل موت لی الا 
رنجد: ری بی ستو ا سک اکھودنا مسلرانوں کے ببت المال سے پا شاہ کے ذے سے کیو کی راگ ی کی مقع سانو ں لوی 
گی لاا سکی موی بھی اک برواجب ہوگی اورکھدائی یش قران اور ج کا محر فکیا جا ن ےگا ہک شاور ص رقا تک > کیو ہے 
را کا کن ے ج بکہ پپہلاحوادغات کے لیے ہے پچ رر ببیت المال میس با نہ وتو گام النام سکی مسج تکی احیاء کے لیے امام 
لرکو ںکواس کےکھودنے بیو رر ےگاء اس لی ےک گام بات خوداسے اما میس دے کے اور اہی یے ار کے ان حطر مر 
نل نے فر مایا ” اگ ہیں اپنے حال رچ وڈ دیا جاۓ و تم لوک انی اولا دک وز ڈالو گے جا ہم ابام کیا کے لیے ای لوگو کو 
نگا لگا جوا کی طا فت رکتا ہواورکھودنے والو ںکا غر چان ماللداروں پ مقر کر ےگا جو بذ ات خودا یکی طاطت میس رک _ 
پا کر ی کم رواتا ن رلکالنا_ مؤ نة شتت ٠‏ افراجات۔ انو ائب 4 حادخات۔ میاسیر احا ب حیثیت» بالدار۔ 

@ قال الزیلعی فی نصب الرایۃء غریب ۲۰۵/۸. 
ر 7 سےکعدرواگی جائییں: 

صورت ستل ہے ےکیشہرو ںکی اقام شس ےکی سی ووض ر چو کی کی کموک ت ہواورا کا پا ہنڈارے کے تت ول تہ 
ہوا موا تمر کیا امام اسمین کےڈے ےپ اا ےی کت کرو سادانوں کے میت الما ل ٹس جوقرارخ اور ج ےکی رتم موا سم 
سے ہرک یکعدائ یککراۓ اوراس میس پان گرا لہ ان ون کے مفاد کے بے ا ےگچھوڑ دے اور اہر ےک جب اس نہر کرای 
اورا پالی ملمائو ںکی منفعت کے لے موک و ا یکا صرفہ وغیروجھی ای کے مال یس سے واجب ہوگاءاس لیے ا یکا رنہ یت 
الیک ور انگ امت گر لئار تا گر E AO‏ 


لے برق ` نو ںکیآپاوکاری کان کا 
نال صقرا کن ےلپزااسے عام امین کے مفادکی ماع یں استما ل کیا ہا ےگ ہاش جاو رارج کا مہ چوک حوادث ومصا کے 
اورای سی رور یات کے لیے رکھا جا تا ہے اس لیے ہر یکعدائی اک عد کے غر چ سے کرای جات ۓگیا۔ 
فان لم یمن الخ فرماتے ہی کر اکر میت المال میس رکم نہ ہوتذ انارو عا کی تیا ط امام ودای کی سے ہرکھودواۓ اوراکیں 
0 0 رو یک ۱ 
افا عامہ کے ےکوی میں اھا ہیں گےہ ہاں جب امام یں اا کم د ےکر اس بور ہوگا تچ رو ولو کہ ال اور پھاوڑا 
بالیس گے ا کی ط رح کے کی وا سخ کے تعلقی حطر عم رھ نے عوام سے فررایاتھاکہ مو تر کتم لبعدم أو لاد کم شی اگ ہیں 
اپ حال پر جچھوڑدیا جاۓ اور حت مام اورحفغا کت وغیرہ کم زور وز یروک ےکوی کا م کرای جاۓ تو پچ رم لوگ 
ایک دن اس تج بے جا چو سک ےک اول دکی بقا یکوک فا کد وت ہار یج مکی ںآ ےک اورم لوگ ایس بناش رو )کرد کے ۔ 
ال !ما مسلمین لوگو ںکوا یکام کے لے جو رک ےگااووام یس جولو ضبرکھودنے کے لاکن ہیں گے یں ا کم 
ب ما مورک ےگا اور جو رام طلب اور لکول ہو کے ان کے ذ سے ماف رہ نکا لقہ اورخر مقر کر ےگاء اور یی اد میس جولوک 
تال کے تقایل ہوتے ہیں ایس قاذ پربیچا جانا ہے اور جو لو کیل جاتے ان ب رکا رر کا لق واج بکیا جانا ہے ای طرح ای میں 
بھی جو کھورے کے لا ,ہوگا اس برکھودنے والو ںکا فقو اجب ہوگا- 
را الان ريه على هله لاعلی بیت الْمَالِء ٤ن‏ احق لهم وَالمَتفَعَة تعد ليْهِمْ عَلّى الْحصُوٴص 
حلص ومن ابی ھم بجر على ریہ فما لر العام وَمُو صر بقبة الشُرگاوء وَضَرَر الاب 
حاص وَبْقَابلَه عرض فلا عاض به» ووراد ان بِحَصرّه حِبَْة اَنَاتِ فيه صر عام عرق الأرَاضِي 
رفسا الربق بَْبر الاب و ا قل لال رمرم بخلافِ الکری لد تملوم. ۱ 
ترنجد: ری نبرل دوسرک یت ا لک یکعدائی ای کے ائل کے ذسے ے» کہ میت امال پہ سے SEE‏ ے اور 
معت کی ای کی طرف لون ے نال اور ناس طور پر اوران یل سے جوا کا رک ے اس ےکی دای کے لیے ہجو کیا جات ےگا تک ضرر 
عا ماودو رکیا جا کے اورض رر عا مم بیش رکا ءکاضرر ے٢‏ اورمح رک ضر خائ سے اورا کے متائل کوش کی ہے لبا ص رر خا کی سے ضررعام 
کا موارض یں ہوگا_ 
اوراگ چٹ جانے کے خوف سے اام یتہر نے اسے مہو رک ےکااراد وکیا اور( ایا ہک ہے سے ) ضرر عام ہو یی زمیتوں 
کا ڈوبنا اور را کاخراب ہون تو مگ رکو کیو کیا جا ۓگاء اور اکر ضرر عام نہ موتو مجبو ری سکیا جات کا یرگ ىہ ام رموہوم ہے 
برخلا فگھودنے کے اس لی ےک ووامرمعلوم ہب ۱ 
اللَاتُ: 
اتعو د )اونا ے۔ ابی ) انا رکرے۔ فحضنوۂ پچ ا سکو چ دریں۔ یف ة ہہ فرش اند یشہ۔ انبعات 4 


و انال جلر(م) 704ھ زین ںکیآپاوکارکی بے اام 


یاف کا رسناءگسل جانا۔ 


دوسرک یک می خریں: 

صورت مل یہ کن رکی دور کیا“ ین EE‏ 1 کھدائی ای توم اور 
الک سی کے زے ہوگیء بیت الما وای سے چوس لامو »یوک جب تہ رکا فا دہ ای لوگو ںکو گا اور ا یکی منفعت میں 
مرف دی لوگ جھے دارہوں گے ظاہر کا لک یکعدائیبھی ای لوگوں کے ذے موی ۔ یھی وج ےک ہاگراب تی یش ےکوئی 
شی سکھدائی سے اک رکرا ہے اسے اکا م پرجبورکیا جا ےک کیرک ال کے حصہ نہ لی مم ابل صن یکا ضر ہے توضررعام ہے اور 
ا کےکعدائی شیک ہونے پوصرف ا کا ضر ہےکہاسے دو نے او رحنت صر فک نا وکا ےکر پوئ ال ضر کے مقا لے میس 
ےون ن پان کا حص ہل دبا ے جب ہک ضر رھام کے ما بے می کو وش یں ہےہ ا یی ضرد عام کے سما نے ا کا ضرر 
نا ہوگااورا ےکعدائی شش شرک کے رید رکیا جا ےگا۔ 

وان اراد الخ ان کا عاص٥ل‏ بے ےک کراب تی نے افقاقی راۓ سے شور کیا اک نہر کےکنارو ںکوخوب موی اور 
بقع بادیاجاۓے ‏ ورت بارش اود ہا ڑآ نے پرکناروٹوٹ جا ےگا جس ےزم بھی او ہو ںگی نع بھی ب باد موی اوررا سے بھی 
قراب ہوچا یک 9۰,7 ۔ اب اگ رکوئ یفص پت کاری مس نیس لگا 
فا بھی مجبو رکیا جات ےگا کن بای ونت سے جب بارش اور باڑھ سے نہ رک ےکمنارو کا چنا نی ہو ورنہ اکر صرف وتم اور 
اند یش ےکی بنیاد اا “تی پخ رکاری ی تا مین کیا جا گا ءکیوککہ یہاں عت 
موہوم سے اورامرموہوم کے تاق نکی سکیا جاجا۔ اس کے برخلاف نہ ر یکعدائی کا ستل س ےکور کی رائی یکی منفعت معلوم 
اور سق ہے اس لیے اس سلسلے میس جج کیا جا ےگا 

رای کے وضو وو و 


7 ا اللَّاِكٔ وَھُو الحا مِنْ کل وجو گرب على أمْله ما بت َم َْلَ بجر ابی ما في الاي وَقيلَ 
اودرو و رود و 


يبرن کل واج من الضررين حاص وبمك ده عَنهُم بالُجُوُع على الآبي با انوا فيه ِذَا گان 


4 4 


بامر لقَاضِي فاسترت الْجَنتانء بخلاف ب ماتقدم. 
تھا : بہرعال تیسر یم اور دہ برطرع سے نائ ہتذ ا لک یکعدائی نل کے ال کے ڈمے ہوگی ا و لکی وچ سے جوم 
با نکر گے یں ء پچ رکہامگ کہا فک رک نے وا وکو رکیا چان ےگا کے دوریم میس ہے اوردوسراقول ہے ےک جر کیا جات ےگا 
ای لے :ون ضز رشن ت را ایک اص ے اوسر رج کر کے اس ضر روان سے دو رک مک ن بھی ہے اس مال کے سک لے جس 
جراھوں نے غ کا سے فی اض گم سے اٹول ہاب باہو ظا ف ال مورت ےج لذ ری۔ 
اللَات: 

لآ ہی ب گرا رک نے والا ۔ ولا جنستان ہچ دونوں اطرافء دونوں جاب۔ 


(EEA SORA SORO i 
ْ ۱ ری یاخروں اک کھدائی:‎ 
فرماتے ہی ںک ہرک تس اض دہ ے جوم بھی جوا کا بای تیم شر و مواور ووی نا وم اور جما عت کے لیے موا‎ 
کم مہ سک اس نہر یکحدائ یک تام تر و سے دای اس کے ال لی سے ہوگی کےا کا فا دہ او رف بھی ھی لوگو ںکو ٹل ےگا۔‎ 
ساح ب یکناب نے معابینا سے اک طرف اشا ہکیاے۔ اب اگ را نراو ماع م میس سےکوئ ننس ا سک یکعدائی ویر ہک‎ 
مر موتو اس کے تخل ددقول ہیں:(ا) ا ی مر پر بچ رکیا چا ےگ جس طر شک انی کس رک وکی رای میس شک کر نے پر بت کیا جائے‎ 
گا وتک یہاں مگ رکا ضر ری خا ہے اور اس کے ویک رش رکا ضررکھی ناس ہے اورصورت ستل میں ا ضررکااز ال بھی ہوککتا ہے‎ 
ای اک دیکرشرکاء نے یدای می جورم صر فک ہواگرافھوں نے شی اور ایر کے م اود ا کی اجازت سے بی کا مکیا ہو‎ 
چک جوم مر ےآ ووو ای سے وسو لکرس اوراس پکھدائی میں رت کے ھ نے سے بج رشکریں۔ اب حطر کی رای یش‎ 
شک تک رنے پ فرح وکا ای ط رع اس سے صو ل کے کی دی خر موک لہا چڑاے ار ےکا چ ےہ اھر ے دونوں سور‎ 
برا ہیں۔ اس کے برضلا ف دوس رکاش مٹش چون جرک کے معام اوراص می ںیم ہے انس لیے و ہاں ہج رکیا جات گا۔‎ 
اجر لق الشفة كُمَ إِذا امتعوْ جَميعًا.‎ 
تر چه: اور پے ت نکی دجرے ر ہوگا جیا ا صورت ٹس جب تا مادگ رک ہا س ۔‎ 
۱ اللغاث:‎ 
وإشفة )پان صول_‎ 
ال]:‎ 


متلہ یہ ھک اک کی تمر کے تنا مم اال ان سک یکعدائی سے کر ہا یں اورا ام س ےرک ہا یں فو ھر ہی والوں سےا کی 
وج سے ان ب برک ہوگا یرتک یہال رک کے پ فمائص کے متنا لے میس عا لوو کا ضر ہوگاءاس چ بت کی سکیا جا ےکا کیوکگے 
نا کے لے عا مکوجیو ریس جات ضا ہے س کہ إذا اجتمع مفسدتان روعی أعظمھما ضررا بارتکاب أخفھماٴن 
ج ب کی متلہییش ووضر ر وما تو ان یس ے اخ فکواخقیا رکیا جانا ت 


7 ور ت دو د سے - 2 کے جو و و و ک9ا و اخ ر ہے دو ۴ مس 3ل( >7 ۱ 
ومونة رې النهر المشترك عَليْهم مِنْ اَعْلاه فاد جاور أزض رجل رقع نه رها عَنْ بی حي ا 

: 2 27 ےو و ے د ےدک 1 سے ص 7 رجہ در ي6‎ Ge 
وفالا هي عليهم جميعا عن اولہ إلى آخره بحصص الشرب والارضین لان إضاجب الاعلى خَفا في‎ 
دہ ا 7ے وے ر ےد 2 و د ر‎ LE ہے 07 برنےءو٤ه وئ۔‎ 
لسُقَلِلاحُْيَاجم إلى تسيل ما قضل من المَاءِ یه وله أن الْقَصّة من الكرى الانِقَا ع بالسُفي وقد عَصَلَ‎ 

7 د ا ہے بد ریا بے ےم ص سے 9 ۔ گی سےے۔ ک٠‏ ص ت د 
لِصاجب الاعلی فلا يَلرََة اِنفاع غَیرٍہء ولیس عَلی ضَاجپ الْمَسیّلٍ ِمَارتة گمّا ذا گان لَه ميل على 

0 92 دلوت و 


ا 7ھ م کا وو کے م2 9٤‏ سے ای 
غیرہ کیف وانه یمکنة دفع المَاءِ عن ارضه بسَذہ من اعلاه. 


QETE ORR OF + i yg 
تتجہ: او رشت رک نر کھوو ےکا صرف جے داروں بے( مشت رک )نہ کے اوی ری کے سے ہوگا۔ پھر ج کی رای کی کی زان‎ 
ےآ کے بڑھ ہا ےو اس ےصرفہاٹھالیا جا ےگ اور یم امام ال وعنیقہ وو کے یہاں ے حط رات صا نین بجا نے ہی نک‎ 
شرب اورزمینوں کے حساب سے از اول تا آخر ان سب پرصرفہوگاءکونکہاوپہ وا لٹ ےکا یچ دا ل ےکی ز ین یل تن ہے اس ےک‎ 
چئے ہوتے پاٹ یکو پان ےکی ا ےضردرت ہے۔حخرت امام ابوحفیقہ وپ کی وکل بی ےکن رکھودن ےکا متقصدسی را یکاٹٹعخ ےل‎ 
کرناے اوراویر وا ےکوی حاصل ہو کا ہے لپنراائس پر دوسر ےکونتح انا لاز میں ہے اورسسیل دانے سیل کی یر لان مس‎ 
ہے جی اہج بک دوسر ےک ست پرا کی سیل ہوہاو کور صا حب سیل اس پت رکرسکناہے ج بکہادیرے پان رو کر‎ 
اس کے لیے !بنیز من سے پا ہانمکن ہے۔‎ 

اللغاث: ۱ 
لإمؤ نة اغاہاتء مشقت ۔ اإتسییل 4 بہانا۔ إفضل 4 زاکہ ہوء فالتھ و۔ وإسقی ہہ پل سے را بکرنا۔ 
لإسطح چت سد چ روکتاء پانرعنا_ 

مشتر کن مر یکعدائی: 

صو رست ستل ہے ے کش رک م کیا ان تا ملوگوں شر :کو نکااس کے کے گن جب کعدا یی از 
مین سےآ کے بے جاۓ تو امام ام ول کے تج ےکعدرائی آگے یھ جاۓ ان سب کے کے ےھر 
ساط ہوجا ےگا حط رات صا تدان موتا ر ہے ہی ںکہ حت ش رکا ء ہیں ان سب بان کے صستص کے بیقر راز اول جا آ خرصرف واجب 
ہوگا اورک یکا بھی صرف سای ہوگا۔ اس ل ےک جھ بای زائد ہوگا اسے بہانا پڑ ےگا اود چوکہ پالی یی ےکا راستہ اور نا لی ال وا لے 
کی زین میس ہے اس لے ایی وا ےکوی دا ل ےکی ایا رع ہے اور جب ایک امرش پان بہانے ٹیس صاحب ای صاحب ال 
کان ہل کر ظا ہر ےککی دا کے اس کے کے ےآ کے ہڑ ھت کے بعر اس سے صصرف سا فی ہوگا۔ 

۱ ححفرت ابام م ول کی کل ىہ س ےکن کھود ن ےکا قعص ر اسل کنیا وخ رکا فا دہ اص لکرنا ہے اور چوک صاحب ای 
کن میں بی مقصد حامصل ہو کا ہےء اس لیے اس پہ دوسرےکولٹع ینا ضردری نہیں ہے اس لیے اس پردوسروں سے نی میس 
جانے وا یکعدا یکا صر واچ ب کیل ہوگا_ 

70 ی ن ای و و ہا سے صاحب اتی کے سے ہو بای ک ےگنر رنے اور 
سس ےک واک صا ف رسا جاب ہے ےکرصاحب ای کے اط سے پاٹ مہا کی ضرور یکی ہے؛ دوہ اپنے اوی دا کی 
زین مٹس جو پالی مکل کی چ ہواسے بندکردے اور برای من سے پاٹ یکو بشادےہ اور ال وا ےکی زی نکو استعال میں نہ 
لا سے ء ای یش بل وا ل ےکی زین صاحب ائ کی سیل ہونے سے اس بے میہلازممنی لآ کرد ال سیل پ شارت منوا ے نی 
ا کی چختدکاریکراے ؛ کے اکر یڑ د کی ھت پردوسر ےکی سیل مولو ساح سیل پر بڑد یک جس تکی ممت ویر ہکا ےکا 
کوٹ یی نہیں ہے ۔کیوکہاسی کے لیے اد ی سے تی رکو بن رکر کے اپنے ےکا انی تیال کن ے۔ 


e AGL DIR ای ہلا‎ 2 


مرح ابر رج ڈ3 ار ۔ہڈ5 8 ہے 3 


الله 
ٿم انما برقع عَنهإِذَا جَارَر ر رص گُمَا د گرتاء وَفیْل ! اد جاور َة هر وهو مروي ڪن محمد كمي 
در ئوہ و EL‏ : 


َال اصن اق له رايا في ااذ الْفَوَمَة من أَهَلاه وَاسْقَله. 
تچ : پر ےار سے اس وقت مرف ا شالا جا ے گاج بکعدائی ا لکی زین ےآ کے بڑھ جاۓ جج اکم نے بیا نکیااور 
ایک قول ہے س کہ ج بکحدائی ا کیہ رک دہانے سے تاو ہوجاے تو صرفہاٹھایا جا ےگا اور یما مھ وش سے مر دی ہے یکن 
oli le,‏ ےکیوکہ مصے دا رگوش رکے او یراو یچ دا نکھو ےکا کن ن 
اللغات: 
لیر فع( اٹھالیا جا ۓےگا۔ جاوز زر ہاسے ورگ جاے ۔ طلفو ہچ داد 

ا و ی کہا ں کک کی را کا خی دےگا؟ 

فراتے ہیں کرقول متت راو ر تن کے معان امام صا حب یہ جو صھے دار سے رف صرفہاٹھانے کے تقائل ہیں ا کی عد یہ 
ےک ج بکعدائی زین س ےآ گے بڑڑھی تب صصرفنہ ٹ ےگا اور ج بتک ز مین کے اا لے می کرای جار رہ ےگا اس وق تک 
صرذواجب ر ےک ۔ ا سے میں اما مہ بھی سے ایک ردایت ردک ےک ج بک جے رارک نہ کے دہانے ا ا 
بڑھ جا ےو ای سے صرفہاٹھالیا جات ےگا کن روات مرجوح ے اورقول اول ی حت اورا ے کوک جیے دار کے ےا کے 
گی نہر کے اوی اور سے دولوں مہ د پات اور ٹا یکا مضراوردپانہکھول کا کن ہےء لپا گر دہ نہ ر سے لے ہوئۓ ہے جییسے کے بک 
او پردانہ بناۓ لو را ما مھ وای ے مر وی روابیت کے مطااتی ا کا صرفو ں تم ہوجاۓ کا حاالگہ ےدرس تال ہے اں لیے 
لو ری ز شن کوا تایا صرف حدق ر ارذ تادر ت ت 


رر جس سلپ و ی کو رڑےهے۔ رر دےےر گدے جو وھ ر س 
دا جاور الگری اَرْضَه حتى سط مَونتة قبل له أن يح الْمَاءَ لَسقى أرَصَه لإنيهاء الگرٰی في حَقهء وَقبْل 
یس له ذلك عَالمْ 2 شرگاوة تفا لاخیصَاصه وَلیْسَ علی آهل الشُقَة من الگری شىء نهم 
ہرود ور ر 


لایحصونَء و لام ابا غ. 
تنجد: پھر ج بکعدائی ا کی ز مین سے تھاو کی یہا ںک کا یکی مخت سا قط موی تو ایک قول ہے ےک انی زی کے 
کے لے اسے پاٹ یکھو نی کان ہےء اس ل کرای کے بی می سکعدائ یتم ہویجگی ہے۔ اور ووسر قول ہے سک ج بک اس کے شرکاء 
فا را ہو جائیں اسے بین نہیں ےکا انتا کی ہوجاۓ اور ہے والوں پرکھرائی سے چچجڑیں اجب ہے یوک 
دہ بے تار میں۱ اوراس کو ہا ہیں- 
اللغاث: 

کری )مورا [مؤنة 4 شقت [اخراج )ت ([شفقة) إن پیا طڑلامحصون چ ووی غار ش 


1 2022 جلر(م) کہ کے سے ےھ یا ریو ںکیآ پا دای کے اام ) 
ںآ ے۔ 
الین]: 

سورت ستل ہے س ےک اکر کی ھے دا رکی ز جن سےکھدائی آگے بڑھ جا ادرال س ےکعدائ یی ذعت اور صرق سم تا 
ہو جائے اب کی اس کے لیے اتی مھ نکوسرا بک رن کات ے؟ فو اس سیل میس دوقول ہیں : 

)اش سکواپی زین نے کان ے کہا کان م کیرات ہی ہے۔ 

(۴) دوس اقول ىہ س کہ ج بکک سار ےش رک ءکھدرائی سے فار نہ موا یں اس وت تک ا ے جال مرن کا یں 
وکا وگ گرا نک رضت سے چیب اسے دیدیا ہاے تاتا امہ سے ا شش ہو لازم ےگا“ چو درس یں ے۔ 
اس یی ش رکا ءکی فراخخت سے پیل ا سے ہیاک یکا نیس ہوگا۔ 

ولیس على الخ اکا ءال یو وھ اب میں ش یک یس ہیں اورصرف پان ہے میں ا نکی شر اکت 
ہے ان پرکدائی لازم سے وک وہ ےار یں اور راع کی ہیں ج بک کوت اورسرنے کا وجوب مرف اورصر ف ین 
اورو ا لوکوں ر ہوا ےہ ان او ری مم دودلوگوں پل ہوتا- فقط والله أعلم وعلمه اتم 


88 


0 اکا جلر(م) BERL DIOR‏ ا0ل اھ وہ 


فصل فالغو ى وَالِخْتِلافِ وَالتَصَاُفِ فِيّْه 


شا رہز ا و ا د 


ظاہر ےک جس طرش بک خوت شی ہو سے ای رخ اس می ڈوئی اوراختلا ف کی تین ہوا سلپ امال شر بک 
بیا نر نے کے بع وگو اوراختلاف کے مقامات اوران سے چا تکی راک چا چارجی ے۔ 


کی د وو سر سب3 


يمح دَغوّی الشُرْبٍ بير اض ! اسَتحسَاناء نه قد يمك بدن الأرضٍ رئ وقد يع ار وببقى 


رو ي 


الشرب له وهر مُرغوب فيه فيص فيه الذعُواى. 
تھی : اورز ین کے خر( گن )شر ہکا ووی اشا م ےکوی یھی ز مین کے اخ ربطورمی رات شر لوک موتا سے اورانسان 
ی زی نکوف روش تکرد تا ہے اور اپے شرب باق رکتتا ہے اورشرب کے تاق رفب کی مون ابا ا کاو یراج کے 
اللَاتُ: 
ارت راث 

زین کے اخ ر ربکا کی : 

ور ست یہ ےک الگ کیش ز می کو چو زک مر ف شرب یں حص ہآ بک وکو یکر ےت سک وی از رو کے اسان 
درست اورقا ب توچ ےکن تاس کے اختبار سے ےکوی 0 یں سے کوک زین کے ارب ابل تحای کبس ZF st‏ 
تحلیک ےکم ہو ا کا وکو یکر کی نس سے پت ایی یں ے بین ین اتات اس برح ت کا خی اد گیا ے 
اورا کی دج س کی کی ز مین کے فی کی شر بپھلوک ہوا تا ےش کو اش ۱ بی ز کا ہرد وسر ےلوک ے اور انی شر بک 
بے ور ا ی ای واھ ا خرن ا طاہ ےضورٹث ث اور وب لہ دوفو ں صرق شرب کے ما تک موں کے ای 
رن٠‏ و انی م7 قدا لیکن ا سکاشرب اپے لے رکا سے اورا ےک فر وخ تکرتا تو ظاہرہ ےک و ہآ وی یتین ا کا 
الک سے اورا تپا شر بکا دو یکر درست ے۔ا اکرکو کرم ےا ا کا وی متا ہا ےگا ۔ 


ب ے 97 ر ر .2و ہو رر و کم رو ر وو د کو گت کے 
وَإِذَا گان هر لجل يجري في اض عير قارا صَاجبُ الذَرْض أن لایجری النهر في ارضه ترك على 


LSTA DEGLI SE O الہ‎ 7 


وعو 43ے ۰ 9۶وس اھ جا وو ورد س د ےو 
خالہء لا 4 مُسْتعْمل لها جْرَاء ائه مد اوخلا بَکُون الول وء قن لم کن في دہ ولم يكن جرب 
علي نة أن هدا التهر له أو اه قد گان ت له مَجْرَاة في هذا النّهر سوق إلى ازم لیس يى له 


مو گر ص 


رلته بالج یلگا له او ار حَقَا مُسْتََقَ فيه وَعَلى هدا لمَصَبٌٔ في تهر أو على مَطٌح أو الميرَابُ 
أَوالْمَمُعٰی فی دار غَیْرہ فحكم الإاخَتلافِ فيا تیر ذ في الشرب . 

تھا : اور جب کی نہ دور ےکی ز مین میس ہہ رد یکن صاب ارش نے پاپ اکا یکی ز مین می نہر پت نب کو 
ال کے عال وڈ دیا جا ےک ؛کیونکہ ساح ب نم رنہ کے پا یکو چاو یکر کے اے استھا لک نے والا سے :نر اتلاف کے وقت ای ٠‏ 
کا تول مت ہوگا پچ راگ رخ راس کے قیے میس نہ داد نہ بی جارئی ہو مگ پر ال با تک بین کن لازم م ےکہ برا یک ے یا 
اس ا شر پال ہار رن کان تھا جیسے دہ انی زین نے کے لے لے جاتۓےگگاءاہنرا ای کے لے مرکا فیس کر دی جات ےگا 
یندا نے ول کے ذد یھر ابی کیت باک وا وا 

ا چت اا کے ا و یس اختلا ف »م 
شرب مس اختلا فک قمر ے۔ 
اللغاث: 

رر ری بر ت ۔ ڈاھیزاب 4 
نال ڈڈمصغلی ہہ پیدرل لک بل 
زین سے دوسر ےکی ی کور وکتا: 
مورت متلہ مہ ےک اگ ریش سکیا خبرہواوردودوسر ےکی زین ٹیش بپ ری ہو یچ رصاحب ار ای زین سے نہر بے 
در ےن اک مکیاہے؟ فر ہے ہی ںکہ ا کی دومھھیں ہیں: 

)وون رصاح ب ضر کے نے میس ہو پا خر ارک ہو ان دونو ں صورتڑں میس اسے اس کے مال بر چھوڑ دیا جا ےکن 
دوب رجو لک تو ارک ر ےگ اورصاحب ان کا اخترائض ییا ہوگاء اس کو گی ختوا یک سک جا ۓےگی وتک صاح ب نھ رکا ا بے 
قایس ہونا یا اس تہ رکا ہار وتا ال کے صا حب نہ رک موک ہو ےکی وکل ہے۔ 

(۴) اود اگ دوخ چا رک ت ہواورنہ یا صاحب طبر کے ای رقاب ہو ےکی علامت ہو چا رصاحبیضجر کہا جات ےک 
بعال تم بین کر کے بی غاب تک کہ پیش ر می یلوک سے یا کے فلا کی زین سے انیقی وغیرہسیرا بر ن ےکی نکی لے 
جال ےک ن تھاہ چنا نارود اسے ار تکرد تا ےا بھی ای ےکن یس مب رکا ی کیا جات ےگا کیت ای نے ابی کلیس تکو بینہ کے 
ذد اھٹا ب تکردیا سے لکن اکر ود ہیں جن رکا و کر ری علی شی صاح ب ایل ےگ نےکر ای ےت میں فیصہکیا جائے 
٤ء‏ لوگ ضا ي ےک البنیة على المدعی والیمین على من نكر 


و نب جلر(٣) BEERS SPIER‏ یئاہت 
وعلی ہذا الخ فرماتے ہی کا یحم پر یصو رت بھی ں: 
() ایی نے وو یکیلک فا کی ضرم کے پا ہا ےکا ہے۔ 
)٣(‏ افلا ںک چت بے کے پان بن اتن ے۔ 
(۳) بافطاں کے پرنا ے سے کے پال گرا ےکن ہے۔ 
(r)‏ افلالیٰ کےگھ میس می راراستہ ہو ان تام صورتڑں می اہ ہے چ زی چا ری سارک مو لکی یا ان بد یکا ظا ہرگ 
زم ہوگا تو ای کے میں فصل ہوگا ورت اے اشبات بالبی ہکا مکلف بنایا جا ۓگا جی یاک انل وا نے سے می سک ایا ے۔ 


e 99 9‏ کے 3 و دے 


اذا کان نهر بین قوم واختصموا في الشرب كان الشرب بينهم على قدر اراضيهم لان المقصود 
الإنتفًاع بسَقيها فَقَدر بقذرہ بخلافِ الطریقء لن المَقصرة البق وهو في اذا الوَاسَِعَة وَالصضَیِقَة 
7 و 7 ب 9 9 پر ا د 3 دع دا ےد رط 2 ےط لړ .ےر 9 و ج5 
على مط واج قن گان الّغلی مِم يشرب حتى مَسْکر اهر لم كن له ذلك لما فيه مِنْ ابال حَق 
و رلک عرب بص ون تَرَاھُزا علی أن بسر غل اهر حتی برب پیم آواطعلځزا 
2 کو ردیتے_ 2۶2۔ ?وو ٹڈ وے ےےر ی روود ا ے رور و ںرے صو ہرد سے 
لی ان يسر کل رَجُل مِنهُم في نوه جار لن الْحَق لهم إلا آنه إا تَمَکنَ مِنْ ذلك باح لَايَسْگر بِمَا 
رس ۶ وو و آکری ر 7رك 9 
ینکبس به النهر من غير تراض لگونه اضرارا بهم . 
رچه: اور ج بگوگی نہ رای یق م کے د رمیا نش رک ہواورشرب میں وو س نلیا فو ان کے مین ا نکی زمنوں کے بر 
شرب ہوگا یوت( شر بک ) مقص د ز می نکی جنائی کا تفار ہے ءابذابق راتفا مق ر موگا۔ برخلاف رامت ےکیوکہ ای سے راستہ 
پیا فصو رہوتا ہے اورراستہ بنا اکشادہ اورک دونو نکر وں ٹیل ایک می رز یر ہوتا سے بی گان میں سے او والا (اپٹی ز کو ) 
یراب شہکرےاورنم رٹل بن اد ےا اسے بی نیل ہوگا ؛کیونکہ ال میں دوسروں کے کا ابطال ہے یکن دہ اپنے صح ےکوسبراب 
کر ےک( سی بن لگا ۓ !خر ) پچ اکر دوسر ےش رکا واس جات برای ہو ای ںکمراد پر وال اپنے حص را بکمرتے وقت ضر میں بن لگا 
لے یااس پر اتفا ق کر سک ایی ہار ٹس ہرکوئی بند کال کر ےکا ہے جاک سے یوت بین اکا سا کے بن کے بے 
درت مونو ش رکا ءکی رضامت دی کے برای یز سے ندنہلگاۓ شس سے ریف جائے ء اس ل کاک سے ای ضر چک ۔ 
لإ اختصمو ا وہ رار ی _ ف انعفا ع پچ فان داٹھانا۔ إضیقة نگ فطانصط پیاطرز ربت ایسکر 4 برک 
نے۔ فڑلو حتت ۔ یکس ہہ یف جاۓ بد ہو ہائے۔ 
۔ ۰ ee‏ 4 م 

ور ا کے ۰۲ - 8+9 چندلوکوں کے درمیا نش رک ہو اورش رکا ءآ ب کے تا ق٦‏ بیس میں ڑ کسان 


7 اا (EET CARI DTC‏ 
کے درمیان ا نکی زمیتوں کے حاب سے شر بک فص کیا جا ےکا کوت شر بکا مقصدز می نکی سب ی کاٹ اٹھانا ےلپ کی 
زین یش جقنا ای گ ےگا ای کے مطابی اس کن یں شر بکافیصلہکیا جات گا۔اس کے برخلاف اگ رات ےکی مق رار میں ڑا ہو 
و یجول ککم ادرک راس کا وگو یکر اور پھر لوگ زیادہ رات کا مھا کر میں نو و پا لکھ راورز ان اور راہ بنانا ے اور ال مقصر 
ی تی اورکشرادہ دولو ںگھ روا نیش رک یں اتا را سے جو رلک اع وکر و پت رت ہے س ےک راک کے مطایقی فص 
کم ردیاجائۓ۔ 

فان کان الاعلیٰ الخ فرماتے ہی کم کے رکا ءاور ےراروں ل چو سب سے او مواگر وون یرش باکر ا سے سے 
کوناننا چا چا انی سکرسکتا می اسے اس با کا ککیس موک کیو ایی اکر نے سے کیرش رک ع کن کا الال ہے اس لی سے 
جات کہ اضر بد کے این ورا بسکمرے۔ 

فان تراضوا الخ ال یکا مال ہہ ےک ہاگ ر سار ے شرا ء اس بات م رای ہہوجا ںیک اد ےو الاش یک بتر لک رانا حصہ 
کت ے زوم ان اتان یں کموک ا ری س 6 ای ا جک منیا یکر ے تو اس 
مورت ن نی ما اور درت ا کک ر ی ی وج ا کن بب و نے ای بار کر 
ال بی اباحت اور چوا زعودک ہآ سے کا یوت ضابطہ ہے ےک الأصل الاباحة فی الأشیاء ن اشیاء یش اباحت اکل ے۔ 
رمال شرا مکی اجات کے إحد بد لگا ےکی اباحت خابت ہوجات ۓےگی تا م بن لگا نے وا ل ےکو چا ےکا اکر وت اورکگڑ یکایند 
کا پرقادر ہو ا یکا بند کا ےکا کو نے می ںآ انی مو اور یکا بن نہ لان ےکا سے کا لے میس پر تاف اود دشوارئی ہو ہکان 
اگ ی کابت د کے کیشر فن اوررائشی ہوں توکو حر ہیں _ 
ول حدهم ان یکی مِنه تھا أو یتیب عله رى مَاو إل برضَاع اَصخابہء ن فيه كُسْرَ ضِفة اهر 
وشغل وج مُشعَرَا بالْبتَاءِ 7 ١‏ کون رخ لابضر بالنھُر رلا بالمَاءِ ويون مَوْضعَهَا في اَرْضِ 
صَاجبهاء نه تصرف في ملك فيه وَلَاصَرَر في حي عَيْرہء وَمعتی الضرر بالتهر ماه من گر ضفیه» 


مو اس ا رج ل 


بلا انبر عن مر َو گن نعل رلڈیة اكا تر لىی. 

تر چه: اور شرکاء یش ےکی ش ری ککواتھیو ںکی رضامت ری کے !را ضہر سے ن رکھودنے یا اس پہ بین کی کا کان یں 
ہے ؛کیوکہ اس میں تہ رک ےکنار ےکو ڑ اورم رک تچ لکوغرارت کے اتی رخو لکرنالاز مآ جا سے :میا نار اسک بین نیا ہو جوضراور 
انی کے لیے لتصان دہ نہ موا ورای بین ج یکی ہہ اس کے ماک کک زین یس ہو( چا ے ) کوک رای لیت مس تصرف ے 
اور دوسرے کے می ضرریں ہے اور رکونقصان کنیا ےک نی وک ے ا یا نکر گے ںی نہر ک ےکنار ےکا ٹواء اور 
اہ ٰکوقصان پچ نا ہے چک پال ا زوش سے بدلی جا سس ب دہ جاک تھاءاوررہٹ اور بر ین بی کےعم میں ہیں ۔ 


Oe: 101 5‏ جک لی ےہ جیب ا ریو یی ای (EE‏ 
اللغاث: 
یکر ی کور ے۔ در حی کی ۔ کسر پچ ڑن۔ ضف کدارا۔ وسین )ر ےرا سے 
رک کنا راتو ژع: 
ور متلہ یہ س ک نھ ر کے رکا ءٹس ےکس بھی خ ری ککو مع یں ےک وہ اتو ںکی رضامت ہی اور یں اعتار 
میس لیے بی اس نش رک ےلو ضرکھودے یا اس بے پان گی ف کر سے ؛کیونکہ بہکی ورت سی شض وو نے میں مرکا نتصان ے 
کال کا کنار ون ڑنا پا ےگا جج بک دوسرکی ورت تن ین ی نم بکر نے میں یش شر ر ککواپے ذا ماد کے لی ےگھیرن اور 
مخخو لکرم لا زم1 ہے۔اوردوفول صورتیں ورس نیش ہیں ۔ اس لش رکا ءکی رضامت ری ادرا نکی اجازت کے لخر ی کی اک 
کے لیے ای ار ےک اجار تاک ے۔ ۱ 
اہن اک پان چی اک ہک اس کے لگانے سے تتو خہکونتصسان مواور دی پا کومقتصا ن ج ر باہو اور وہ 7 6ے 
وا ےکی ای ذائی زین ٹیس ہو اس صصورت ٹیس ا سے نص بکر نے ۷ھ “0 ےت 
ک یوضر رک یں ےلپ ایر سورت درست موی کیونکہ انسا نکی انی کیت مل ا لکا ہرتصرف درست اور جات ے۔ 
ومعنی الضرر الخ فرماتے ہی سک نم رکھودنے سے خ رکا ضر ونی سے جوم جیا نک کے ہی ںکہ ای سے نہ رک کنا ر لوٹ 
جاۓگاءاورضہرکے پان کا ضر دای طرع ےک بین کی لگانے اورض رکھودنے سے پیل جس تی رفا ری کے ماھ پان ہر پاتا 
کھودنے کے بععداس تز رقا ری کے ساتھ پان تد یچ4- 
والدالییة الخ فرماتے ہی ںک ہنم پر رہٹ اور بس کا ےکا بھی می یم سے مکی اکرش رکا کی رضامت ی جولو چا ے ورنہ 
نیس پاک نقصان دہ نہ ہو ا تد سے اور اکر غم ریا ای کے پالی کے ےھر موتو ہا یں ے۔ 
فائا: دالیة ے رہ کے ہیں ا سکی سورت ہے ہولی ےک ایک بو یککڑکی ےکر ای میس چ نات میں اور پچ راس چ ڑکر 
کک ہیں نس سے پائی باہرآ تا ے سائیة جسے چ ںکہا جات سے ا یکی ورت ہے ےکہاونف ای اور مضبوطا الو کے کل کر 
ا کے ترو یرہ یس ڈول رتا ہے جس ےک بای باہرآ تا ے۔ 


14 ہم IS‏ 
سے سے و ر 


سر ےھ 2د ر و ہے ہت بے 
زی کی کک لزان ور مل تز لا یت از کو ق معن 2ہ ان ينقض 
ذلك يريد ذلك رر يون ذلك لاه صرف فی خالص ملکه وضعا وَرفعا وَلاضرر 
بلق گاء باخذ زيَادَة الْمَاءِ. 


ھن : اورکوئی شیک نے بل کک نہ بناۓ تی ےکی تو مکا اص راس موتا ےہ برغخلاف اس صورت کے ج بای آر یکی 
تا نر واورد ہی قو مکی شی رخائش سے لی ہو پچ رصاحب ترا بے بل بنا اکر اسےمضبو ماک نا جا ےو اسے یقن ہوگاء یا ہر( پیل 


2 آنْا صلی جلررم) بجی ا (OETA‏ 8 
سے ) مقبوط بے تھا اورصا جبنم رن اس فذڑ ناج با اوران سے پالی لیے مس اضا یں ہوگا ت اے تن جوک کیرک ووی 
ولس انی لیت س تر فک رر ہا ے اورزیادہ بای نےکر رکا اواقصا نیس ار ہا سے ۔ 
اللقاتَ: 
طجسر ‏ ہگ إقنطرة بل 

ایک1 د یکاش رک نہر بر بل نانا: 

صورت ستل ہے سےکنہر کے چندشرکاءئیش سے کی ش ری ککو یقن کیل ےک دہ ضبر پہ کی ہزات ےکیونکہ مہ ریس س ب کا 
اشن راک ہوا ہے جیے اگ رکوکی ماس رات چن رک والوں کے درمپان شترک ہو ان یل ےکی کے لی بھی اس راتے بے مل ویره 
تی رک را اسی ط ر کو ھر کنا درس تی ے ہے ی ض کک اش ریک کے لیے یں وخیمرہ مان درس تکیں سے۔ 

یں کے برغلا ف ارک ی قش نمی قو مک فص خھرسے رال رگ بد داد دو ای شب ری بل با چا ہے یائں 4 
پل سے بنا ہوا واورود ا ےآ ڑا چاہتا ہو E Ea‏ ء۷ E‏ 
وو El RT‏ 
دس اتی کلیت می لی بنانے اور نے کے توانے سے قر کر کال اتارک کے 


۔ إیستو تق 4 پخت/رنا_ 


روگ و ادھرہ۔ کو سرش و ہج ما وق کو و ا سو و سط کے ا 

و ی وو ری و ار سک ہت کي 
۱ او بالگویٰ وکا ا8 اراد ان غ يوخرَمَا عن فم التهر يجعلا في اربَعَة افرع مِنهلاحِبَاس الْمَاء فيه 
EE ES‏ لن 


ہرس کے 


قِسْمَة الا في الصْلِ يعجار عة الکو رصقا من غَیْر عار اسف والترفع هو اة لم کن ق 


زچه: اود اسے تہ رکا من کنا کر سے سے کیا جات ےگا اس سل ےک و ہن رکا کتا رمت د ےکا اور بای لے بیس اس ےن کی 
مقدار ب اضاقہگرد ےگا اور ایی تی جب مورک کے زر لی مارو ہو اور ای رح جب مور یکوضہر کے من سے کے جانا چا سے اور 
اسے نہر کے منہ سے جار اھ ےکنا چا چ( تو کی کیا جا ےگا )اس سل ےک ای یس لی رک کاپان کادخول بڈے جا گاء 
E‏ نس انی موری کو یچ او ےک نے کا اراد ھکر ےئ 32 تول کے مطابق اسے یقن ہوگا اس ل ےک 
املا پا نی کیم مور کک یکنشادگی اود ا یکی ۶+ ساد یکا اتبا سی بی عمادت ہے ایا ای میں مو 
قم تک تبد ٹینیس ہوگی۔ 


ہے و 


اللغات : 


فم ا د پات یکسر الو ڑ دے_ خلا ضفة ب کارا ۔ کو ی پچ وکیا مورک ن رکاذ کی دماند۔ 


و انال SE O2‏ جاک للا ھتہ 
رکا دباشکشاددکرنا: ہکشمادکرنا: 
ہت ا عبارت می تیر و میم ے تل نکی سے مان سی کے میں 
(۱) پہلا ستل ہے ےک ہاگ رکوئ ینف یرک من ہکشاد ہک رن چاے س ھت کیا جا گا وہای کر نے 
یں دولتصان ے۔ 
(۴) ر کنر لوٹ جا گا۔ 
اور اش ےکن میں ی کی مقدار بڑھ جا ۓگ او ج بش کہ میں ایک تصان برداش کیو سکیا جات نو بع 
دوفتصا کے برداشت کے ا a‏ 
دوصرا سل یہ سے ہاگ رش رکا کے ورمیان مو ری اور ای کے ذ ر ای یڑ ارہ ہوا مول اس صورت س کی 2 وای نای 
شاد وک رکا تی یں ہوا نکاس بھی درک روز کان 
تیر اسل ہے ےکا رکو انی مور ونر سے ار ات بی ےکرنا چا ہے نو بھی اسے اکا ن یس ہوک ا 
مس ھی جو کے اند پان کے وک اھ تر زی کے سادا کے حت می پال دال جوک او چرس ےکسا سے دوسرے شرکاء 
و 9 ۔ ا کے برغلا اکرکو ت ابق موریی اور :ا یکوادی یا جےکرنا جات ا کو بین 
ایی ا ی ون یق ن کے راشا 
غی سکرر ہا ہے لپا ای سے دتو مون عقت می سکوئی تی بی مورک ہے اور تی کی ش ری ےک قصان جور ا ہے اس لیے اس اھ کی 
ارتب 
٠ ۲‏ لقَسمَة وَقَعَّبُ بالگ ئ قاراد اَحَدهَم ان يقم بالایام لیْسَ له الك لن الْقَِيْمَ يرك على و مہ 
تنچہ: کن رت a‏ 
لی کہ برای چیم نی ھا ہر ہو ےکی دجرسے اسے ا یکی قد امت چو ڑ دیا جانا ے۔ 


اللغاث: 
اینا: 


پچاکوی پا مدکھا tc‏ 


صورت ستل یہ ےک ہاگ ایک ھجب ش رکا خر کے درمیان نالیویں ےق ینہ کی یم موی مو ادد برش رک کے کے میں 
مور ی انور نای کے رجہ انی کیم جاری مو پروی شریک ا شیم وت مک کے نوں کے ذر یی مکرنا پا ے اس طور کہ ایک 
شیک پور سے دن ہے پان نے اوردوس اش یک دوسرے پور ے دن انی لے اس ش ری ککوای ار ےکا اوراخمیارکیس ہوگاء 


1 آناہال بل LOE DIOR‏ زینو ں ابا وکا ری کےا 
اس ل ےک زات شم میں جو چ روات ہوٹی ےا کوا یکی قد امت پہ پاق رکھا ہا ا ے اور ای سے پیٹ ربچھا کی جا ۔ 
راوگان کل نهم گیا مُسَماة في تهر حاص ليس واج أن برب وه و ِن گان صر بل لن 
لرگ حَاصّةء پنخلافِ ما إِذا گات الگوی في النهر لغم و ِكل منم ان ي هرا بن اء 
گان لَه ان يري في الگویٰ بالطریق الاولٰی. 
ھا : نبنا می تا شرکاء کے سے کن موریاں ہو کسی کے لیے مورکی با ےکا ےہاک روہ اس کے 
ای کے سل ےرت رمال تہ ہو ال ل ہک ریت مان ے۔ برخلاف اس صورت کے چب مور مال م گی ہر شس ہوں »یرگ ہر 
ش ری ونم ام سے ابتداء نود ےکن ہے لپ ااا کے مود یاں بڑھا ےکا درج اون ہوگا۔ 
شہرسے اج راس کو ہٹانا: | 

مورت متلہ یہ سک اگوی نہر ری نای فو م اور جماعت کے درمیا نش رک ہواوداس تہ ری ہرش ریک کے ےنیس 
موری ہوقو ا بک بھی ش ری ککو بین نیس س ےک رودا کی مور یکو اورکشاد ہک نے یا رمک مور یکا ضا ہک ےک اوی وی اور 
اضاف درش راء کے لے اقصان دہ بد با د ہو بر سورت اضا کرم ا ن ہے وتک کور ہش میس ان سب کی رک رک 
اک ہے اورش رک اک میں شرکا مکی اجازت کے فی تر فک نا چائنییں سے ۔ اس لیے صصورتت ستل می لک کی کی شیک کے لے 
سرک ہنا اتی موی مورکی میں اض فکرن چا رکیل ے۔ 

بخلاف الخ اس کے برخلاف کشت رک نہ رتاس ہو ب خی رضم موو اس میس سے ہر ہرش رکیک کے لی مورک بات اور 
بی ہوٹی مور میس اضا فہک تا دوٹوں چ زی درست اور ہا تد ہی کیت جب نھ راشم یس سے ابنداء ہش بک کے لیت یی بی 
چیرکھودن چائز ےلو یمور یک یکیا اقات سے یذ بد رجہ اولی ہا موی _ 


ہیئے۔ گ۔ و لاو ہے کو ٤د۔ودے‏ ےھ ا نپ 7ھ ۰ وق 91 
ولیس لاحل من الشرکاع في الٹھرِ ان َسوق شربَة إلى ارض لە اخرٰی لیس لھا في ذلك شرب لان إِذا 
م پر دو مدھے ود 


ا ت ھا ر سرب >> 7001 ,2 o‏ ر ںہ 2 

تقادم العهد یستدل به على انه حقه» وکا ذا اراد ان سوق شربه في ارضه الاولی تی یَنتھیَ إلى هذه 
2و 2 کی رومی ےگ ر وو a‏ اص ق ےر 7ے وص کو ےو 
الارض الاخرى» لانہ یستوفی زيادة على حقه اذ الارض الاولی تنشف بعض المَاء قبل ان یسقی 
لد ITE‏ و ھراعر نے گے کے ووو ٤و‏ ےہر 9 س ا ے 3 رر گے ماوق ر2 
الاخریء وهو نظیر طریق مشترل اذا اراد اَحَدهم آن یتح فی ابا إلی دار اخرای سا تھا عَیُْ سان هد 
الذًار الي مَفمَحُھَا في هدا الطريق. 

چه: اور شرکاۓ نہر سے یکویھی بی نننیس ےک دہ اپنے شر بکوای دوسرکی ز من ش لے جاۓ جس ٹیس انس کے 
سل شرب نہ ہو وتک جب ز بات تہ مم ہوجا ےگا او وہ اس کے ذد ب اتد لا لک ےک کے ہا لکا O‏ ہے اور ا ہے بی ج ہک 


72 اا TORO:‏ ا کےا یڑ زیو ںکیآ با راک کا کاع جا 
شف نے انی ککی ز مین شی انشرب نے جانا پاب کہ دہ ا یکی اس زم نک کک جاۓ وہ وہ ا ےن ےی دہ( ی )ضول 
"ےگا ءال لی ےک بی زین دور کو را بک نے سے سے کے ا بذ بکر ےک اود ینرک راس کشر ہے ج بک 
اس می کوک شر 000 چا سے اورا کین ا گے کک sonl‏ واوا رت 
نے 
اللغاث: 
طیسوق ہ چلاۓےء نے جاۓ -تقاد م کل ہواء برانا ہوا پڈایستوف یصو لکرے_ ؛لاتدۂ بت بن بل تج 

رک نہرے خرمتعلقہ ز می نکوسی را بکرنا: 

ضور سل ہے س ےک اکر ری ون و رفا یھی سے کی کی ریف کے لی یتین ےک دنا 
شرب اٹ کا اکا ۲ن ل لے جا جہاں شرب ناوراک نہر سے ا ذم ن کو تاق رہ کیک اکر اسے بیافقار دید یا 
E O E a A‏ اور شر ب کی مرا تن 
ےک رک ہرس ملا داشر ب می ران س کو لک ای کے دوشرب ہیں عالاکک اعرد تراک کے فلاف ہے۔ اس لیے یھی 
ش ری ککوکوئی ییا کا مک ےکی اجاز نین دک جا ےکی جس میس دیگرشرکا کا صان ہو یادہ چیر نوفا دک سبب ہے ۔ 

وکذا الخ ES SG‏ یت رن ان 
رت ا IE‏ الزن کے شرب سے اتتا ای لے جانا ا کرای سے دوس کی ی سکوی را پر کے ڑا ے ہک 
میں سے یئ می در ےیٹرکا کا ضر ےہا ےک ایا E‏ سے زیادہ یی وضصو ل کر نے والا ہوگاء 
یو ہیی زش نکچ پان چ بکر نے کے بعد یآگے پان با ےکی ادرائں حوانے ےا کاپان دوسروں کے پان سے زد 
ہوگاء اور ظاہر ‏ ےک تن سے زیادہ بای لے یں دومرو ںکا نتصان سے اورشرکاء یش ےکی کیش ری کے لے نقصاں چان ا 
صان د ہکا مک رنا درس یں ے_ 

وهو نظیر الخ را ے ہی کہ ال جس یا نںکردو ست زر ران شر کک اطھ ر ےج کا امل ہے ےک ہگ رکوئی راس چتد 
لوگوں کے ورمیا نش کک ادان ن ی وک رن کن زوا ر یش ر ہت واو ر دور ےآوا ی ت ےکرابیہ بد ے رکھا ہو 
اورا یں راس ایک ی مون ط لی شت رک میں راستہ ہو اب اگر دوش ریک یی چا ےک دوسر ےگ می ایک 
درواز وگول ے اورا کا راست کی ط ران شت رک ے ملاد ےا اس بین ن یں ہوگا کیو ایی اک کے ےط ران شت رک کے رکا کی 
تخراد بڑھ جات ۓےگی اود ای کرای دارھی ای راو شنررک کے راتی وھا یں کے بس سے دیرخ رکا مورد لزن ہوگاء اک طرح 
صورریی ستل میں کی لی شر بی ککو بیان کل س ےکہدہ زنر کک شرب سے اپنی امک فز می کراب شہکرے ہج کا شرب ال فر 


کے ا 


ابی رل2 ےھ ردو گر دوج رد سے ہر 


۱ و أ5 لی بن لیکن فی ار لاص وین گری يته أن َس بب ڈو 


OLS BOŞE O_O أ‎ 

گے سر جچ سید E‏ عو کو ا تق ۔‫ ر سم ا ر ٤د‏ ا 7 ھور رت ر دور 

ارضه کی لائنزء لیس له ذلك لما فيو مِنّ الضرر بالاخرء وأكذا إذا اراد ان يقم الشرب مَناصفة بیٹھھا 

کے 2 م س 2 گے ت 2 ےکس ص کچ س اس ر 1 ص 2 دہ 3 2 

لق القسْمَة بالگویٔ تَقَذمَتْ إلا أن یََرَاضَیاء لن الح لَهْمَا وَبَعْد الترَاضیٰ لصاجب الأسفل أن ينق 
2 


پاپ سرک کے ر2 2 ر ا ڑگ و ب ور ت و سو 7 8 
5 ه : 2 7 ۰ 7 7 


زچه: ادراگ رخ رخمائص کے دوشریکوں یس سے اوبر وا لے شر یک نے م ماپ 7ن ا RS‏ ےی 
مورک یکو ہن دکرد ےتا کہا ی کی زین سے پا بہدجائے اور ش ننمناک تہ ہو ا ے شیا کی ہے کیک اس ل دوصر ےک ضرر 
ہے اورا ہے بی جب ای نے ہے چاپا کشر بکوآدھا آ دعا ہا ت لی کیرک پیل کی مور لوں سے مڈ ارہ ہو چکا ے۔ الا ےک دولوں 
شیک اس پررائشی ہو چا ہیں »یوک دونو کا ن ہے اود ریضا من ی کے بعد ہے د ےکوی س ےکا ری مکش کرد ے اورا ییے بی 
ال کے بحعداس کے ورٹا ولوک بیو ہے »کوت ی اعارا شرب سے اک لی کشر ب کے سا توشر ب کا تبادل مکنا گی ہے۔ 

ویس بن دکردے۔ طلفیض 4 بان ہا لاپ کت ۔ و مناصفۃ ک1 دھا7 رما 
دو ےںش ریک کے ماپی کا راستہ بن دکرنا: 

Ty‏ راص یس دول وک شر بی ہوں اوران کے درمیان چندموریاں شک ہول اپ ان دولوں 
یس نے اوی دالا ریک اکر اس متصد ےلو مورک بن کنا پا ہے اکا کی زم سے یاف ہہ جا اورز ین نمناک نہ ہوا ا سے 
یقن اوراحقیارکیش ہوگا یرتک ایا کے یں دور ےک نقصان سے اورا ںکی زین کے س وک اور پا کے !خر ہا کا خرش 
ساوک کک شیک کے لے دوکر ےاونتصان چان ےکات نہیں ہے۔ 

۵ 00ر ناکر ے ر72 
727 ا دن ایک شریک لی نے اور پان دن دوسراش ریک بان ےا یکی درست نیس ے او ری ش ری ککوا کر نے 
انیس ے یوک تیم اآکوی مدرم ے اورمقدرم می اگ رکوئی خرالی کی کا متصمان تہ ہو پر بلاوجراس می ترسم درس ت یں 
ہےءہاں اکر دوس راش ری کبھی اس پرراضی ہاور دوگ قم بالمناصفہ (ن فنص یکر نے بے ) آمادہ ہو کوک حر نی ہے کیو ای 
دونو ںا ے راس بده ری اور تار ہوں کے سی کے مطاب کل درآیر ہوگا تن اس رضامت ہک اور بب ارے کے بع ری 
صاح ب اف لکو یران ہوگاکہ دو جب پا ے ا شی موت کر کے شیم پا کو یکا مطالیہکر سے کیرک شرب می قم پا ناص درتیقت 
شرب کک شر بکاتبادلہ ہے اور ادل شرب گل سے اپا اسے اعارا شرب مانا گیا ے اوراعارہ ٹل ما کک اور صاح ت کو 
مر ونت لن رتا ےکن انا تی A E‏ شی اص کے کا با کک ہوگا اور ای کے بح دای 
کے ورنا ھی ن لے گا۔ 


و قڈٹےر F۶‏ ر 


الِب مما يورت ريوط بالإنيفاع بعييه» بخلافي الع وَالّهَة وَالصَدَأة وَالْومِيَة بذك يعن بهذا 


۶ اہی جرح وص OER‏ تع 


الود عَْتَ تجوز لمرد ا َالو لِم اوه لیس بَالِ موم تی لَاَصْمَنْ دا قى من شرب 
غَيْروء ودا بَطلّتِ اعود قَالوَصِيَة بالل باطل, ودا ليلح مُسَمّى في الْگاج حَتى يَجبَ مَهْرُ لعل 
پر رہ رت ےہ وَلَاتَصْلْحُبَدلَ الصُلُح عَنِ الذّعُراىء 
۱ ا i!‏ بشیء من ن الْعقود, 

تنجد: اورشرب ان چچیزوں یش سے ے ج راث ٹن ہیں اور اس کے کین سے اتا کی وعیس کی ہا ےہ برخلاف تق 
ہبراورصصدقہ کے اورا فقو رک وعیت کے چنا چ تو د ہا رکس ہیں یتو چہالم تک وج سے یا غر رکی وچ ے یا ال دجس ےک یہ ال 
قوم یں ےتیک اکر کی نے دوسر ےکی شرب سے کبیا یرک فو وہ ضا یں ہوگا اور جب مق دی پاطل ہیں تو پھر لکی 
وی یکرم بھی گل ہے۔ نج زشرب؛ لاح شی ل مہ بن ےکی صلاضی تگچھ یمیس رکا یہا لک کک م کی واجب ہوتا سے اور نکی شرب 
ول ٹن ےکی صلاحت رکھتا ے یہا یال ی کرت پر تعکر دہ مب رکولوٹانا واجب ہے ال لی کہ جہاات فا ی سے اورشرب دکوئی 
پر رہ ش4 


رھش 
تما شرب میس دراشت وہہ کے اکا 2 

مور کد ی سک شرب یٹ وراشم کی چا رک موق نے اوران شرب سے استتفذا دک ےکی وسیک یکی جاسلتی ے۔ 
کون قرب مورت اورم یکا کن اوران کی لیت ہے اجس رب ا سکیا 120 جر جا 
یں ای بی اس کیت شرب میں بھی بیدونوں چز سیسات 

اہن شر بکو ی ا یداد ردق ہک ےکی وصیت جاتر یں ے چنا نیرکوی اس طرح وی تکرنا کے ان ا کین 
وا فک ارا سر نت ال ےو کن من ات سی ی 
دزن کے بی شر بک نقد ارمعلو م یں ہوگی اور یہا تیل اور ون یں ہے اس لے ےہول سے یا ا لج کرای ٹیس ووک ے 
ك 7 
تقوم او یلو ککیں ہوتاء اس لیے ان حوالوں سے ا کی تن ال ہے اور جب ت گل ےن ان چیہ ںکی وی“ یو ںکر پا 
وی کار سب کہ بیگھ باشل ہوگی۔ ال ےہ صا ف سیر بات ے الو صیة بالباطل باطل جن ال2 اروک .ول زی 
وع تکرنابھی اگل ے۔ 

صاخب پرایے نے شرب کے مال توم د ہون ےکی تلت یہ میا نکیا ےک اگ رکو یف 7 0 
را ب کرد ےا اس برغا نکیل واجب ہوتا الاک اکر شرب مال قوم ہوحا ر ن ران واجب ہبوت انس لی ےکی 


9 آكامے جررھ جک ڈیو رت ےجیک ای reê‏ مارک سض 

شرب می تقو مکا نہ مون ی وا مور اے اور یتقو مکی بی درست کد سلپ اا کا ہرد یر دی درست کم ہوک اور نہ تی ای 
اموراو رتو وک وی تکرنا درست ہوگا- 

٠‏ وکذاالخ ا 270 )٢؟۰۲٣پٹ۷|ه!ہٰ‏ ٰٰ۷'۷سٰ) 
مرش واجب ہوگایاعورت نے شرب کےعو ل کی و اس ن شرب کےعو تو مب کی صلیم داجب موی ۔ ای طرب اگ نی نے 
کی ووی شر بکو برل غلع قراردیا نے کی درس تی ہے اور ل ہ وی ج بک مر یکا وکو برستورقائم اور برقرارر ےگا 
ان سب امور کے عدم جوا زی رمل ہے ےک یمر برل فح اور ول کا مال قوم موتا ضرو ری ہے اوشرب مال یں ے با ار 
مال ےت بچھراس میقم ی کدں ہے اس لیے دو ضرف مہرب تا ہے ی برل قلع اور د تی بد یح اور پھر شر ملو کک یں 
موتا ای لیے اس جوانے سےبھی ا سے ہروغیمردہنانا درس ت نیل ہے ءادرا کی عق ورو بھی پابندکی ہے۔ 
لياع اقرب في دی صَاجبه بعد موه بون اض گُمَا في حال حَاته كيف يصع الامَام؟ لمح ان 
يضم إلى رض لَاشِرْبَ لَه يهُا بان صَاجبها م نكر إلى قيْمَة الأرْض مَع لشب وَبدُْنہ قيرف 
لفارت إلى قَضَاء الذِينِء وان لم جد ذلك اشتّری على ترک اميت ضا بير شرب نم يضم القِرْبَ 
الا وَباعَهُمَا صرف ال الى تمَي الٌرضِ وَالمَاضلٌ إلى قضَاء ايء وَِذًا قى الرَجُلَ رص ار 
مَحَرَمَا مَاءٗ آي مها فَسَال مِنْ مَارهَا ذ في اَرْض رج رها َو رت رض جاره يِنْ هدا لاء لم يك عليه 


سپ و دو ور .3 او وو 


صان لانه غیر متعد فيه . واللهاعلم. 
ر : اور لک شر بک موت کے بعداس کے قر میس زین 7ہج ج7 کیا جا گا ججیہاکہا یکی زی 
میس ایی کد ںکیا جا سلتا اور امام ( قر ض ہکا )کی اک ےگا؟ تو ام یے س ہک ای شر بکوالیکی زین سے لاد ےکا شرب تہ ہو پر 
ا کک ز ش۲ نکی اجاژت سے ز ن اورشرب دوفو ںکوفروخ یکر و ے پچ رارش مح الشرب اور ار پرون الشر بک تیتوں یں غور 
کر ے اور فرق ہواے ادا ا صر فکرے۔ اورا رم بی ز ین نہ الو میت کے کہ سے شرب کے بی را ایک 
زی خر نے اک مم ریک لا لے ادر دلا داپ کی کی ای م۲ رک سے اور چول ہداے قفا ےکی 
و ر 

اور جب کی نے ای ز شی نک ورا ب کیا ی ای می پا کرو ا کین اکا پا دوسر ےکی ز کن ٹیل ب گیا اورا ےڈ بود اس 
لی سے اس کے پڑ کی زم ننم موی تز جج دانے پا ںکا ا یں واجب بوک ای لی ےک وہ اس میں تعر یکر نے والایں 
ے۔ واش ام 
اللَات: 

E Es‏ 2 - نزت 74 موی 


a. 


77 اہ جلڑھا Tu KOLA DAIR‏ کےا اج 
مفلس مت روض قر شک ادا جگی کے لی شر بکی کع: 

ال سے پیل ہے با تآ چ ےکہز می نک وچھو زک ر رف شر بکی نل ق چات ےاوردی ا یکا ہر اورصق درست ے 
اک شر e‏ اک یش نس پر تر ہو اوراکی عالت می اا یکی موت ہوجائے اورشرب کے علاوہ 
ادات دی ن کاکوئی زرد موتو ا کا تر کے اداکیا جا ےگا؟ فرماتے می ںکا یکا شرب ل فر وخی نکیا جا گا إاں امام ۱ 
وای ین کے ےد یڈ بل ور تر می سے کے پا سے ای رکا ے٠‏ ۱ 

.0( ععزرت ی ی کک ا ا ا 
ان لکی اچا زت سے ز ن اور شرب دونو ںکوفر وخر کرد ے ال کے بعد تما بکر کے درک ےک ار مع الش رب اور ار بدون 
الثر بک تیتوں می ںکیا نفادت ہے چاچ اکر اش مع الشر بک تست ایک رار ہو اور ایش بدوان الشر بکی تمت ساو ہو 
ال تمت سے ات وما حب ارت لکود ید ےاور ای تین سو( ٣٠١‏ ) می کا قر او اکر ے _ 

۱ (۴) دو ری صورت مکی صورت کے بیس ہے جن کا مکی یہ ہ کر امام وقت میت سے کہ یہکوئی ایی ز ین خر برے 
ہس کا شرب نہ ہو اور بمرت کے شر بکواسل ز میلع سے مل اکر وولو ںکوفروشتدکردے اس کے بعد جوز یا نکی تر بار یکا کرڑہووں 
صاحب اش لکودیدے اور ج باق سے اسے میت کے قر مکی اوا کی ہل صر فک ےہ مددوط ری ہیں ان یل ے جس رای 
ہوا سے ایا رکر کے میت کے مر تقر کابو جا ارا ہا ف ےگا رصرف ال کے شر بکوفروش کیل كیا جات ےگا ) 

واذا سقی الخ ا کا حائل یہ ہے اگ ری ٹیش نے اپ بای اہی زم نکوسیرابکیا یا اس شی پا کروی اور کرس 
زان سے پال رای کر کے دورس ےکی زین چلاگیا اور ا خر قکردیایا ا یکی فص لکوقان اوی تو جم ٹس نے اتی 
زی نکی ہےاس پرکوئی ضا نٹ ہوگا کیو ضا ننحلم اور تحد یکر نے پر واجب ہوتا 2 ےلو 
تعدب یں ہے اس س کہ اس نے ایی زین یس تمر کیا ے۔ ہاں أ اکچ والے نے دو سر ےکی بای شی اہو ا سے سے 
سے زی دہ پان س کک ہو راس سورت میس اش شان داجب ہوگا کال رت می اک طرف ھ0 
9 ء0 


ىَ 


444, 


) نال جلڑگا LAFE DIOR‏ نے وای اشیاء سے بیان یں  _‏ 


سناب پے ایشا 0 0 


چھ 2 


: ل سے ربا‎ ٦ 

سای شرب کے بع دکتاب الاشر ہک ہیا نکر ےکی وجہیے س ےک دولوں بی اختقاقی کے جوائے سے مناسبت سے بای مج 
لت اور اترپ دولوں ”ی س اا تن پیل اور شرب حاکن یں گر 827 شس صرف مالک ان > 
ج بکاش ریش نف رکا کی بیان ہے جوقرام ہے اس لیے پیک شر بک یا نکی گی لود اب اشک بین ف مد ہے ہیں ۔ 

اشرب کےا ام وسال جیا نک نے کے لیے صاحب پرا نے باب کے با ےکا بکاعنوان قا مایا ہے :جس سے اس 
بات کا پد چنا کاک چا کاب میں ہے ہی کے تاق مسائل بیان کے کے ہی گر جنگ یما یکی ر ہیں اوران کے احکام 
کی ایک دوسرے سے الک اود چا یں ای لے لف کاب سے منواان تق مرن ےک یتوائش ہے۔ 


سي بها وَھيَ جُمْع شراب ِا فيو من بيان ځُکوټا. 
تڑچه: اکتا بک اشر ہرک گیا ھا لائک ہو دشرا بک جع ہ ےکیوکہ انس یس اغ ہے اکا مکابیان ہے۔ 
لاعت 
اکتا بک واش رہہ کے نام سے موسو مک تن ےکی وجییا کے ہو ئے امام ید ورک فرماتے تو یت 
احا م وسال بیان کے گے ہیں ای لیے اس ےکتاب الا رہہ کے ام سے موسو مک د گیا ہے۔ 


ل الأشربة سی ربعا لمر وهي و الب اذا غلا واشت قدت بالرَبد» رَالعَصِيْرٌ إا طبع 


کو ے ہے 


8تت كل ين رَه لاء اكور في الجايع الشَوْر وتقيع التمَر وهو السكر وٌلقیع 


7 نال جلر(م) EOE SIOR‏ یھ دای اشیا سے بیان جیا ۹ 


َي إِذا اشد وَعَا . 


تی اج فرماتے ہی سک را مکی موی شرائیں چار ہیں (ا) تمراور وہ اگو رکا شیرہ ہے جب جو مارے تج ز ہو جا اور اگ 
یکن گے (۴) او راو رکا شر وجب اسے اتا یھدیا جا ےکا کے دوقھائی سے ہوسا ادد ددی طلاء ہے جو ہا صن میں 
ور ہے( ۳دث ورے(م )شج ز نیب ے جب دہ یز ہوک رج مارنے گے۔ 
اللَات: 
ظاخمر 4 | اگوری 2 رآ طاقذف لزید اگ م ہو جاے۔ فالغلیان 4 جو مان مرو و 
ہوجانا۔ مإ ن‌قیع مشیر شریت۔ 
چا رتا رالو ںکا بیان: 

اعجارت مل شرا بکی پا ہیں با نکی یں جن یش سے پوس کانا تم ہم ر یکیقیت اور مات ,یقت بی ہے 
کہ جب او رکا شیرہ جو مارنے گے اورخوب تی ہوک راگ مار نے گے اوراس میں نش پیا ہو جا ۓ ے ویر بن جال نک 
بنا رام ے۔ 

دوسرکی کم انور کے ای شی ر وکیا سے سے اتا ز ادم ای جاۓے ےکا کے دوتھائی یل سے ۹۵ء فص رصت ہوجاۓ اورصرف 
۵ ند باق ر ےا۷ مہ بیز نے جامح مغر اس یکو طلا کے نام سے جیاننکیاے۔ 

ر شرا بک ری م خر سے نی نی بیس کیو پارے ڈا لک بچھوڑ سے ہا یں اور پکاۓ یھی اس میس جو او رما E‏ 
بیدا ہوجاۓ ہہک کی رمت میس داشل اورا کا پیا ی ترام ے۔ : 

چوک ی میب ہے ا کی تقیقت ہے ےک بای س مش ؤا لکا ےے وفوںک تک چھوڑ وی ہا ےک ای می نثراو رت زی 
بیدا ہجاۓے اورا سے ہے دالا انان از ن کو شتے شرا بک کل پا ہیں ہیں ج ومنو الاستعال ہیں اورا کا بنا ۶ا م ے۔ 


ساس ے۔ 


آا الْحَمْر قالكلام فيه في عَشَرَة مَوَاضِعَ مَحْدُھا في بيان ہر می مت 


وهلا عندنا وهو المَعرُوْفُ عن اهي اة وهل العم + قال تعض الَاسِ هو اسم لکل مشک تر © 


سی تو ا REE 99~ E:‏ 


عليه السّلام کل مسكر خم ق9 عَليہ الم" م الْحَمْرُ مِنْ مَاتینِ الشَجرتینِ وسار الى الْكَرَمَة 
َالحَلة وَل‌نَه مشق من مُحَامَرة لفل وهو مَوجود في كل مُسُکر۔ 
تنجد : ریم رتة اس یل د چ کلام ہے ان یل سے ایک ا لک ماحیت کے بیان کلام ے اور وہ اکور کیا پا سے جب 


کہ ہوجاۓ اور ہے تما سے ہا سے اور کی ایی لقت اور اہل کم کے یہاں محروف ےش لو کھت می یکر رسک رکا نام سے 
او ئن ا ارشاوکرائی سے برض آور چک نا تر ے اور پک ار ناکرا بی ےک نھراان دونوں درضتوں سے سے 


ARRAS 22 ai‏ داش کے اش چ 
اد رآ پل نے اور اور . ر کے ورش کی طرف اشثارہ فرمایاء اورا کرام ےن سے اورت مر 
می مو جوزے۔ 
لالنی کی الک مة اگوی تل اللہ ہجو رکا درشت۔ امخام رة ڈ ہانپ لینا۔ 
رح 
© اخرجہ مسلم فی ڪتاب الاشربۃ باب بيان ان ڪل مسکر خمرء حدیث رقم: ۷۳۔ 
@ اخرجہ مسلم فی کتاب الاشربۃ باب بيان ان جمیع ما ينبذء حدیث رقم: .٠١‏ 
نرےگزقیل ا 

ابی کک امام تہ ورک وی کی تق رر مورت گی ادراب صاحب ہر کی باک ہے چنا چ سے کش رکانامآتے بی ذ جن 
یں د ماگ رذ کے ہیں :جن جس سے سب سے ہی بش نم رکے پان ےق ہے نا اورک کی ال اور ری جب 
راورنشآور ہو جا ۓے ال وقت ای پت رکا اطلاقی مواق رکی ما کا ہے بیان ہمادرے یہاں سے اورا کی سییر وتو تیج اہی لشت 
اورابلیپعلم کے درمیان شہور ومحروف ے_ 

ا ماب الظو ابر ور هک اخلاف: 

ال کے برقلا ف اٹلا اور احا ب خواہ رکا نظریہ ہے ےکہ مرن آور خر سے خواہ وہ انگو رک کیا پاٹی ہو یا یک اور مو ان 
حضرار کی وکل ہے دوعدشیں ہیں- 1 

0 کل مسکر خمر ن ہرنشہآور زر ہے اس حدیث سے وجات رل ل اس طور ہے س ےک ای ںی الا طلاقی مرن 
ڈور نئرقر ارو ل گیا اپا کی ماحی تکوانگور کے با فی کے ساتھ ا لکنا ورس نئیں ہے۔ 

0 دو ریا عا یٹ ے ے الخمر من ہاتین الشجرتین ی ران دوورشزؤں ےش ہے اوآ پ ہا نے انور اور 
وت کی ضرف اشار: ایا اس ےبھی معلوم بوتا ےک رت رکا ہوم و سے اور اسے ما وعنب کے سا تح خائ سک رنا 
ارت ن ےب 

ان راتک وکل ہے کرش ام اقل لین تق لوتر او رمغلوب ہے ےن ے اور شآور :0 
خلب اورصاح پس کو موکرد بقی سے٢‏ اک لیے ال جوانے ےکک مرن آدر چ ز ےرک طلا ہوگا۔ 


A‏ ف ا ي اک کے 1> ہے دے ہے 9 م ° ھت مس 3 دے لس 7 اک 9 (I5‏ ی ود 
ول انه إسم خاص باطباق اهل اللغة فيما ذكرناه ولهذا اشتهر استعمالة فيهء وفي غيره غيرة ولان حرمة 


وا سس ۔ 2.1 7 ر م ر کے یس س وي وی ار 7ے سا ر وکوت و د 
: ب ی نيه شحمره ن یہ 
الخمر قطمیة رهي في عيركا ظنيةء وإنما سمي مرا لتخمر م لالمخامرَته العقل على أن ماد كرتم لايتافي 


CEES 


Ty‏ و N‏ ہے ور ودر ر شوو رور ووو و و د 2 9g‏ ل 
کون الاسم خاص فيه قان النجم مشتق مِن النجوم وَھُو الظھورء ثم هو اسم خاص للنجم المَعروفٍ 


ر آاب OER SYR De‏ ری چ 


الكل مَاظھَرَ رهت کور انيار رَالْحديْثُ لرل ين وي ہی رالتاني ا به بي ن الک 


سے" 


تنج ری دمل ہی س کرای لفت کے اتقات ےراس چک ہم ا ہے کے ام نے یا نکیا ے اک ےا می نر 
کااستعالمشہور ے جج بکراس کے علادہ یس دوسراہے اوراس ل ہک ری ےکی سے ج بک رٹ رکے ملاو سی سے اورٹھر 
کی قو تکی دج سے ا کا نا تم ررکھ امیا ہے نہ اس ک ےم لک پان ےک دج سے علاددازریں جو یم نے جیا نکیا ے دوخ ری نام 
وای ہونے کے متا یں سے چنا چم بوم بت ہے جو غور ےی جس سے بینم ایک مروف سار ےکا اسم خاک سے 
ہک را رہد نے وای چ کا ا درا لکی ہت یتم ری ہیں۔ 

ر وت و e‏ ا کا ا ا کت ات 
کے اکن ے۔ 


اللَاتٌ: 


طاطباق ) اننال [إتخمر 2i‏ پودہوناء اتر ہونا۔ لام حامر ة 4 چچمپالھنا۔ 
مرف تر ھی مت حن ومل: ۱ 

صاح ب وکاب ے یہالں ے مارک دل میا کی سے جس کا اسل ہہ ےک ای اش کا اس بات انقاقی نکر 
جج او رکا 30 ے اور ای ن سق رکا اطلاقی واتعال شہور ہے چنا ماش رای س ےک الخمر ماأسكر من عصیر 
لحب 2 ور ےن ہآ ور ر کا نا تر ہے اوی ہوم ای کے سات ای ے اور اس کے علاوہ کے لیے دوسرے نام ہیں ء خلا 

شی تھمرکے ےی اور ویک رنشآور چ ول کے ل کر وغی روک نام غا ہے۔ 

د ری کد کل یکر کیم متشق ہے اورٹمر کے علاوہ دن کر ا کی می ے اب اکر مغ رر رش رکا اطلاقی 
کرد یں و س بکی حم وی ماننا ےگا جو اصول ش وت کے منائی ے, معلوم ہو اک غر صرف اورصرف عحعی رحب کے سا تد 
ایس ہے۔ 
فر ان القت کے استد لا لک جواب: 

وانما سمی الخ یہاں سے خر یی تال کی تی ری وکلک جواب ےج کا سس شس 
وول کو ستتور او رمغلو اکر سے ات ان کا ا خی ات ر کو کر ات و ۱ 
سب سےذیادونشہآور ہوتا ے ای لے ا یک کھت ہیں ء اور گرم لی بھی 7 واو 0 امت 
ہیں یم اک ہآ پ کچ ہی اذ یی ا کش کے نام ہونے کے متا نہیں ے چنا یھ و یہو ر ےش لیکن یھی 
وه ایک حر وتار ےکا نام سے کہ رطام رہونے والی چ رک٤‏ ای طر ح سور ستل یں اکر نامرو اتل کی قراطلا ہوم - 


(nt OR جم کے مر‎ Û yg 
ےئن دوع رنب بھی کے لیے نمائس ہے۔‎ 

والحدیٹ الخ صاح ب کاب یہاں سے ات ملا "کی اتد لا لکردہ اعادی ٹک جواب دے ہو فرماتے ہی سک ہی 
حدیث کل مسکر خمر کے تلل تار صد یٹ می م ن نے یو ںہ یکیاے لم اجدہ فی شی من کتب الحدیث اور 
رای کہ ھذالیس بغابت من النبی صلی الله عليه وسلم‌اورری دوس کی مث ن الخمر من هاتين الشجرتین لال 
ےھ رک لخت ا کان م اور ای اور وی با نکرن فصو دیس ے بای ےن رکا گم بیا نکر نا قصود ہے اور اس بات کے فو جع مبھی 
قا ہی کا سم جیا نکرنا ہ ےکیون ہآ پ توف کی بعت میا نگم کے لے مو ہے نہک ان اساء ولخات کے ےکوی اس 
سو رود سرت تو 
یی طرح ے۔ 


کر و ا ا ITT EE‏ 2 پل > نے ہے 5 ور کو فا 2 
َالانی فِيحَد توت هذا اسم رَه الذي دَكرَۂ في الکتاب قول آبي خَبیْفَة روب وَعِنْدمَمَا إِذَا اشتد 


220 


ہے ددع ہے وص 9 کاو ےہ ںہ 4 دہ روو ری کے لوہ ی ای رو کرو تا 
صار خمراء ولایشترط القذف بالزبد لان الاسم يغبت بهء وکذا المَعنى المحرم بالإشتداد وهو الموثر 
: 3 ابل Gf‏ ے3 کس ا 
في الفسَادِء ولاہی حنیقة ييه ان الغلیانَ بداية اليْذََ ماله برف الزبد وسکونه د به َير 
لکوت ان واحکام ھ۶ بالنهاية به کَالْحَد راکقار الْمنْمَعَلِ وَحَرمَة لع وَقیل 


ووے ۶ 23 وو 


بوخد في حُرَمَة الشرب بجر الَاشْيداد حيطا 
تنجد: اور دوس الام ای نام کے ثایت ہو ےکی جد کے بیان ل ہے اورت د ورک می ہے ج ہیا نکیا ے وہ امام اب یف ول کا 
قول ہے اورتحفرات صا کین ا کے یہاں جب یز ہوجاے دنم رہو جا ےگا او راگ مارنا شر یں ےہ اس لی ےکہاشد اہی 
ےک رکا نام ٹا ہمت ہو جات ےگا اورا ےکی اشنلد اد ےت امک نے وا ےی بھی خا ہت ہو ایس کے اور بجی فاد می مم شر ے < رت 
اام م وی کی وکل نے ےک جوشس مارنا شد تکی ابتداء ے اورشر تکا اکال اگ مارنے اورای ےت اہو سے سے ہے اس 
لی ےک مج اگ ماد ےی صا فق را ہر ے الک ہو ا ہیں برا انچاء ا کا دار ہوگا گے مد اور 
علا ل من وا ل ےکوکاف رکہنا اور کی حرمت اورک ہانگ اک ایا ط سے آنمگ سرئاو کن 
اللات: 
إالمو ٹر ار اوراعمیت رک دالا۔ ظا لغلیان چ ج مارنا۔ طابلدایة چ ابتراء ڈالقذف بالز بد ) ہاگ کم ہو 
چانا۔ فإ بتمیز پا چرا ٢ر‏ ے۔ الکدر کل پیل گلا ہٹ۔ تاط4 جوڑا چات ہے بار ومٹاط منایا چا ے۔ ا کفار 4 
کی رک نا کا ف رق ارد ینا۔ مسحل پچ علا لے والا۔ 
شرا بکب گی ؟ اما صاحب اور صا یک اخ ف: 
د متقامات شل سے یردورامقام سے کا بیان سک رکش رک ب کہا ہا ےک ؟ اس سے میں امام ام ول کا قول ہے 


و ناب رم ےڈ ہو Li AERA‏ اش 
ےک جب صي ریز ہو جا جاک مارنے گے اور ای بی چو مارنے ےب ا ےن کہا جات ےگا جیا کا سے پل معن 
کیا جا چا ے: حضرات صا ن تا کا نیہ ہے ےک ھاگ مارنا ش رط نیس سے بللہ یے کی عص ر یز ہو جائۓ وور مو ہا ے کی 
بوت اشر اوی ےکم رکا نام خابت ہو جات ے اور اکر کے فوت کے لیے اشر ار کے لاد و کی اور یڑک ضرور یں ے اور 
کت بھی جوت ہوجا تا سے :اذا اشہ ادجی سےکام پل ہا ۓگ و رجا اک ویر مار شر یں مدگا۔ 


امام ساح بک دل: ٠‏ 


کی وی کی وسل ہے ےک جوش مارنا کی اورشر کی ابتراء سے اورشرت می ال وق یکیال اورعروح 
پیراءوزا سے ج ببھاگ ٦‏ جائے اس لے ےک چھا ک٦‏ نے ےن رکےاجڑ ایک دوسرے ےگل پا سے ج میں اور رصا فق رگندگی 
او 0 سے الک اورمتاز مو چان سے ادر وگ اکا مشر ا نی ہوتے میں اورامو رطع می اناپ کا داد ہوا ےا 
ورت ستل میں کی یمر جیت کے لے ا کی انتا کی او رآ خر ی ال کا اختبار موگا اوج کی آخرکی عالت ھاگ مارک ا کا 
کون ہوچانا زاش ر ےکن ادروت کے لی صرف اشتہ ادکائی نہیں سے کہ اشقد اد کے اتی چیا کے بارت بھی ش رط اور 
ضروری ےہ یے شرا یکی عمش ای رکا اقبار ہو جرا رط ہوشی اک کو جاک مار نے واس حمی نو رکو ےک 
تب و ای بعد جاری موی ورندگںش ںای طرحع اگ کوٹ ی ئل مرت ہکی اائی عالت یا کی با تی صورت ت انختیارکر ےگا فو اس بے 
عدداجب ہوگی ور نک امش اکوئ یف رکوعلا لتا سے تذ جب کک دہ ماگ مار نے وا ےممعیر کاک رکوعلا یں کے اس 
وق تکل ا لک یگنر کی جا ۓگ یکیوکلہ بدون ہاگ مار ےرات نیس ہکا ای ط رع خھرکی کے کرام ہونے می بھی بی 
ھاگ مار نے والا یلو تیش رر ےگا او راک ب ررس تک رار ہوگاءلذ اصرف اشتد اد ےتھک ینمی کو اہ تکرنا ورس نیس ہہوگا۔ 

وقیل الخ فر ہا سے ہی کش لوکوں نے شور ہدیا س ےک شراب اکور بی ےکی حرمت میس اطا طا صرف اشحند اد پگ لکر 
لا جا سے اد یوار ادد سی یھگ دی ہآ ےکیش رط ن لی جاے ک ارک زیادہ سے زیاددام اح سے اک ازور 
ا 


ز_ ن کے ر 


وَالثالتُ أن عَيْتَه حرام معلول بالسكر وَلَامَوقوْفَ عَليهِء وَمنَ الاس ءَ مَنْ انر حرْمَة ينها وَقَال ان الشکر 
لھا خر کک ٰ9 9م" 
0 اعت الْحَمر ۶9" 
مِنهہ بخلافِ سَائر الْمَطعوْمًات. 


ھن : ترک بات ےکرک ین ام ےاور در نش کے تھے مول ے اور نہ بی اس موقا ف سے مان لوگوں نے 
ین نرک ع ت کا کیا ہے ادر کا ےک ا یک کرام سے کیو کر ی سے فسادكجا سے ادرو( فاد ) کر اللہ ےر وکنا ے؛ 


رر (rt AERA DITO e eli‏ 
اود ےکر سے ءکیوللہ کاب ال کا انکر ہے اس ل ےک ہکتاب ال نے ف رلو ری ق رار دیا سے اور رکا بی کرام موتا ے ء او رات 
EE‏ ےکآ نے غ رکو را مقر ارد یا ے اور ای پراہضاع عق ہوا ے اورا ےک ی کرک مل ال کے کر 
کا دای ہوتا ہے اور ہے چی شر کے خواص یس سے ہےء ای لیے زیاد و شراب ہے سے شرا یکی لزت مم اضاف موتا سے برظلاف در 
وات کے۔ 

اللغاث: | 

ڑعین چ بز ات خودہ چ ړک اکل او رتقیقت السا ر 2722 بل ڈالنا_ وإ حجو د )ا ارا ار جس ہہ 
اک گی اتر داد )بتر ر بڑھتا ے۔ الاستکٹار ب4ز اد وکرناءمتقدار بڑھانا۔ 


ترک پٹ سن کی ذا تام اورٹس ے: 

ر کے تخل جن ول متقا مات می کلام ہے اان جس سے بیتسرا تقام ےا لکا حاصل یہ ہ ےک اک علاء وفقتہاء کے یہاں 
یں قرام ہے وام وونش ہآ ور ہو یا موی ت کی حرمت اس کے نش ہآ ور ہونے برمعلول اورم قو یں ے١‏ سس کے برغلا فض 
ای شا م اورت د ام بن تون ور ہک ری ہے کی رامک ہے بلک وہ رترام ے جون شرآ ور موسق ان حرا ت کے بیہاں 
میٹ رکا دا کہ ے ے ج پک مار ے ہا رم تق رکا دار ر پراورائں کی بر ہے تدام ین عون وغرەک وش ور 
کرس رکا رک فضاد چ اورضا دا ق کر ے ٹر ےکیں اس لے مت وع ینارد ے با خر ے ۱ 
یں ہوگا۔ 

صاح ب کاب علیہ ال رہ اع لوگوں بے اتی ٹا رای اور ہر یکا اھا کے ہوتے فرماتے می ںکہ لوگ خا بقلت ٹمل 
ہش ہیں انی جات ےک ہی فرصت میں اپنا حقدہ درس تکر ی ںکیونکحی غ رک حم تکا تا کی نہ و کر ہے؛ اس لے ہکم ےکتاب 
اکا ا کار ے کیو کاب اللہ نے ”انما الخمر والمیسر والأنصاب والأزلام رجس“ کے اعلان ےر ریس قرار 
دیا ے اور ر ہکا تل ی ۱7م وتا ےء چنا ایک مو پف رآن نے رمیا ”اولحم خنزیر فانه رجس“ اورفرمان رک رض زیکوک 
2 اردیاے اورف رکا شی نع ام ہے الب اج ہیں رہ ام ےت یی ری حرام موک اورا کی رمت سے اتا راا ر کاب 
کوک زم ہوگا او کاب اول ہکا ہکا رک ر ہے اس کی ق ری مم ت فک رجح یک رہوگا۔ 

وقد جاء ت السنة الخ فرماتے ہی ںک کاب الد کے اتر ات احاد یی مت اتر ہ لت رورا مقر ارو یا گیا سے اورا یکی 
رمت پرام ت کا اہتاع عق ہوگیا ہےء چنا نج صطرتعمردبن عا می ول سے مردکی ہے ”سمعت رسول الله خا یقرل ان 
اللہ تعالی حرم الحمر والمیسر الخ“ اسیط رح فلیہ الت سید نا عثان جن عغان سی اللدعنفر ماتے یں ”سمعت رسول 
الله ا يقول اجتنبوا الخمر فانها ام الخبائٹ“ ان کےعاوہ اور متجرراماد یٹ ہیں جن میں مین ترک یحم وآ ارا 
کیاکی ے اوسر وی ہک یکوئی تریس کا یکئی ےک سے باتک ہہ پلا کل قرام (reel)‏ 

ولانہ قلیلہ الخ حرمت ق ری ی وکل ہے ےک غ رکال اس ےکی رکا دائی موتا سے اور کے سے پٹ ہکا اود ہے سے 


72 اپ RE SSE‏ نے دای شیا ء کے مان شر 
یراب ہوجا ےکی طلب بوق رک ہے اورطلب پرطل بکا بڑھنا ہر یکا اص ہے می وج ےک انان جقنا زیادہ ےگا اسے ای 
میس انی 79۳ ا یر ار رک مقر ٹل پر ہوا اوخ رک مق رار یل اگ ر ران مر رنشہ او رسر ے خالی ۱ 
رق ہےتا م اس عالت شی کی دجترام بی رک ہے نم رکے علادہ دن رکو بات وش رد با کا ستل ےو ان یل یہ با کنل 
سے اور یں بہت زیادہکھا نے ےلذت اور چا ہت و وت ہے ب ا ۹ یا ےکہزیادہکھانا فو راو ری پا 
کررچا ہے۔ 
eee 2‏ بعل رهد 
بيد لته حلاف السنة المشهورة وَتعِلیْلَ لتَعديَة الإسم» وَالتعليل فی ال خگام لافی السْمَاء, 
تنجد: پگ رر مت تم ریس وارد ہونے وای ی جوارے مہا ملول نویس سے اکی لے اعم وی مرا کی طرف تعر یں 
ہوگاءامام شاق ول ا سے ومک مرا تکی طرف تعر یکر تے میں کن مہ مار از امکان سے٢‏ ای لی کہ رسد ی شور ہے فلاف 
ہے اورامام شای ول کی بیا ن کرو ٹیل نام کے متحدی ہو ےکی سے ج بک تقایل ن الا کا معجر ہے تقایل ن الاساء۔ 
اللَاتٌ: 

ڈمعلو لہ" 94 اھ کا برارعلت مر ہو عل والا ہو 0۶ ایک چ سے کا وی للا ۔ ڈڑالتعلیل 4 
مال مو لکرنا کی اعت پ دارم اردینا۔ 
شراور ویر ور سرو پات یں فرتی: 

صو رت کل ہے کہ ار ے مہا ں کی ق رترام سے اور بترم ت کر اور ش٦‏ ور ہو ۓ زا لے کے نی اتر اول کن ے 
ای لے ا سک گم دی کرای کی طرف تعر یکی یں ےیہر کے علاذہ دنگ رار TT‏ 
ےء ابا تیر علو لکومعلو لکی طرف متعد یکر ےکا کوقی سوال نہیں سے اس کے برخلاف امام شای ول ا وا شر ےک مکو رر 
کرات کی طرف تعر یکر کے ان ےکی نیکوگھی مر ام قرار در ے ر پیل ار ا ڑم وھد از امکان ے٢‏ ای لی کہ 
عل یک جذیاد وہ تعر یکر ے ہیں ( تن بنا مرج اقلق لکومغخلوب او رست و رک رن )دو عار صرف اکم کے محمد ہو ےکی ہے 
کہ احا مکی ج بک شر لعت بل اع مک اقتپار ہے اساءاورلفا تکاس ای لیے ا نکی بیا نکر دہ علت ےن رکم ویک کرات 
کے اا مکی طرف تعر یمیس ہوگا۔ 


رالراب بع نها َجسَة يِجَاسَة عليه كالول رتا با بال لال الْقَطعية على ما باه 


ترنجد: پچ بی راہ خی ساوشں سے تاب ای ےیک دک قلیرے جات 
ہے چیم اکم جیا نکر گے ہیں۔ 


ہے وای ا شیا ء کے ان میں 


رآاب RDI De‏ 
تم را ست فاط ے: 

فرماۓ ہہ کشر کے تنعل چوٹی بات یذ ہکن شس رک ےکرٹھرٗس ھاس فاط ے کے شا ب کس ناس فلات ے: 
کوت کی تا ست وای قط سے ایت ے اور ولا لقطعہ ے ایت ہو نے وای اس ت نل موی ہے اس ےن کی نچا کی 
تیاس فلمو 


ہ1 و کسی وی او ووت 4 


والخامس انه یکفر مسحلا لانگاره اللي القطعي. 

تتجہ: یرت ییک ھال کاک باک کک 0 

تخح: TT‏ | 
: ۱ 2ل سر رھ گر سات 7ھ تھا ھت 

وی تی اورت ت نی کا تاب اٹہ ے اکا لمزم نے او راب ایت ریا مک راف ےک زا ا۔ 


رو ورو 


وَالسَادِسْ سوط کیج لضت تنج رَعَاصِبهَا جر يهان الله تعالی لما 
نَجَسَيا فَقَد أَمَاتهاء الوم يشر بورنهاء یر عليه السّلام ان الذي حرم شربها حرم بيغا وال 


س “ا 


تَمَيهَا ء و افوا في سط ماله والاصع انه مالل الب ع تميل الها وَنَضِنٌ بها . 
تنجہ: ی بات سان ےت میں تر کے موم ہو ےکا سو ط ہے بیہا لت کا کو پلا کر نے وانے بر اور ا کوقصپ 
کے وانے پرعا ن یں داجب ہوک اورک بھی ار ہے اس ل ےک الل تھالی روس قر ارد ےکم ا کی فو ا نکر دی 
۱ سے لہا کا توم ہونا اس کے اع زا علاصت ہے ہآ پ نے فر مایا نس ذات نے شراب زاوا قراردیا ہے ای ذات 
E‏ یھی مرا قراردیا ے۔ 

سرت غا چیا ےکرک بات ےا نے م اتتا فک گنی ہک د دای یھی و کی 
TT‏ 
اللغاث: 
قرم يی چک تی ہونا اور وٹیو رکھنا۔ پا معلف کے ضا کر نے والا تآ فکرنے والا ۔ ومیل نہ مال ہوثی ہیں: 
ھان ق ہیں۔ اتی جا ےکی ہیں د سے می ںین لکرلی ہیں۔ 
@ تقدم تخریجہ فی تال المتفرفۃ من البيوع. 


شرب ال اتوم ے؟ ۱ 

A TT TT 
کی سان کی رکو ضا کرد ینا سے یا اسے فص بکر لیا ہے نو اس پر ضا نک واجب ہوک اگرفم روم ہوتا تو خلف اور‎ 
ناب رن امان نہ ہوتے لین یا نکا عام وجب ہہ تتا دبا س کر لدان کے تق میں متتو میں ہ ےکیونلہ مال ستو مکو‎ 
لک اص بک رنے سے عمالن داجب ہو ے۔‎ 

ولایجوز الخ فرماتے ہی کر رکو ہنا اورخر یدن بھی مسلمان کے لے جائ نیس سے وتک ودای ےت رس اور نا پک 
رار ےکر ا لک نی نکی ہے ج بک شر کے اوراس کے تقوم ع ار نک و ے اور یش اید نے ڈ جل ورسوا 
کرد یا س مکون ہوتے ہیں اسےعزت اود متام دی وانے ای لے اللہ کے عیب سرک ر دوعا ماف مات ہی کح ذات 
والا صفات نے تر کے بی ےکوقرام قر ار دیا ے اک ذات اق ےھ کی نج اور ا کا نکھان اوراستعا کر نا بھی ام کیا ہے ء اس 
لیے جس رح شراب ہے سے بچنالا زم ہے اک رح ا کا نک ےون ی کان کے کا بھی ضروری ے۔ 

واختلفوا الخ فرماتے ہی ںک ہما ۓےکرام ن ےنم رکی مالیت کےسقوط اور عر متو کے جوانے سے اختا فکیا ےکا شن 
ارول ا یہ س ےکر ال ہے اور اس کے مال ہو ےکی وکل ىہ ےکا کی طرف لوگو ںکا میلان سے اور اس کے حصو لکی زاطر 
او ککوشاں اور بنا لنظ رآ کے ہیں اورتج رکی ایک ایک بوند کے لے بخالت او رو یکا مظا ہر وکر ے ہیں۔ 


رہ سے ہے لی وکین أن شس ٹا 
مور یہ مم سس ولو گان الین على دی ِن 


3 E 


يو ڈيه من تمن الخمرء لملم الاب يستوفي هن بها فيما بينهم جائز۔ 

ترچه: اورک کیاکسی مسلمان برش ہواورتفری فر کر سے اس ر لواو اکر ےو صلیان کے لیے اکا لین 
عطال چ اور نہ ھ ون کے لیے ا کا دینا علال ہے اس لی کہ میک باط یکا من ہےہ اوریاس کے قضہ میں پا تو قصب ہے یا 
بات ہے ا ںیل کے مطاقی جوفتہا کرام نے اختلا فکیا سے کے مردارکی تق میس او راگ ررش ذئی پر ہو وونھر کےشن سے 
اے ادا ءک رکا سے اورق رخ خواو اران اے کک ےلیو زمیوں کے 820 

اِللغات: 


آوفی چ پرا لرااراکر ریا ا نا[ الاستیفاء چ و را لور اوصو ل کر لین 51ھ“ 


شراب سے مال شر ہ چو ںکا ٠‏ ۱ 
صو رت صل می ےک ہاگ ر +0 رترت ہواوزمت رد ٹر کے سے اس قرف لواد مکنا چا نو درست 


اور ہا یں ےی ا مروا کے لیے دیا از اور تی نر افش خواہ کے لیے دنا جات ے٭ اس ل ہک لدان کے جن ٹیش مال 


9 آل الہاے tt DERA DIES:‏ 
توم میں ہےء او یر پر چون نگ گنی ے او رکی بج بھی پال سے پذرا اکا شس کی ل اورترام ہوگا اورسلمانوں کے لیے ا یکا 
ین دی ناکرا درست کیل ہوگا۔ 
وہو غصب الخ رباتۓ ہی ںکرصورت مہہ قرش کے پاس جیشن ہے ا کی دویشیتیں ہیں۔ 
ابوسعیر برو ویر کے ییہاں ہے مال خصو ب یوت ال نے شرل تک اجازت کے ای راس ب ع کیا ے۔ 
اوراوٹھ یقدادئی دفیرہ کے ییہال بیشن ال کے پاش ابام ے اور تن مال مخصوب ےق رض ادا ءکرنا چات سے اور نہ دی 
ات اران قر ر را وکر ےک کول راک ے۔ 
ات اگ رترخ ۷ی زی پواورڈی سک ر خواءکور 24 ےق رض ادا ءکرنا چا ےآ ہے درست ےکیوککہ ذمیوں کے 
ھال ق رک خر بد وفروخت درست ہہ اودا کی ع چان ےڑا اس وا سے زک ےک میس مر مال قوم ہوگا بے 
تر شک اوا کی درست موی _ 


َالسٌابع مد انف بهار ل 5 لفاغ بالنجس رام و راجب الا جتتاب ب وقي لقاع ب به اقترا 
ر چه: اور سای بغر ے اا کی رمت کوس سے اغا ترام ہے اور اس لی کہ ہے داجب الا چا 

ج ہکا نے ٹھانے ہش اال ےت بت ماک رتا سے۔ 

اللاتٌ: 


لالانتفا ع لاان 0 ۔ الا جتناب پچ بچناء پر زک ناء پہا و یکرنا۔ الا قتر اب قرب جانا۔ 
تنح: 

مت سس تو ےرت اور فدہ اٹھانا درست اور چا :یل 
ہے کیو رف ہے اورٹس سے اتفاغح رام سپا شر ےکی اشقا ام ہوگا دوس ری دل ىہ ےک رآ کرم نے اعلان 
”'فاجتبوا الرجس من الاوٹان“ کی رد ےق ر ے ایقتاب داجب ہے جن کرای سے اٹھانے می اس سے قرہت باش سے 


اس لیے اس جوانے ےکی ترسح شان حرام ے۔ 
وَلَِنْ ان بُح سارب وَان لم َسْگر بَا وله " عَليْہ لسم "من شرب الْحَمٰر قادو فان عاد 
دوروو ۶پ 


َاجِلدوٰه فَاِنْ عاد فاقتلوٰه الا أن حَکُم لمل قد انسح قبقي الْجَلَدُ رعا ِنعَقد اِجْمَاغ 
لصحا رضي الله نهم وَتقْييْرَ مَادَكْزنَاه فی الْحْدُد. 

تر چه: آھدں کٹ بی ےکشراب پنے والے پرعدلگائی جا ۓگ اکر چنشراب سے اسے نشتہآئے اس ےکآ بل 

۱ کاارشاوگرائی ہے جوشراب پییے ا ےکوڑے ماردہ اکر دو بارہ پیے تہ ھراو سے مار کان اگ رتیسری مرج یذ اتک کر دوک ن نک 


9 03 جلر(م) NSCS ILD‏ ہے والی اشیاء کے بیان یکن ۹ 


مذو ہو کا ہے لبڈ اکوڑے کنا مش روم دس گا اود ای بحرا ت یا اع عقر ہوا چ ادر کی مقار وی ہے سے ہم 


تاب ارودخ یا نکر کے ہیں۔ 
اللغاث: 
مید عد گا جاے۔ طالجلدہکوڑے انا۔ ڈانتساح ‏ سو مون ۔کالمرم ہونا۔ إتقدیر ) م رمق کہا 
ےکنا الطبخ چ4 پلان'۔ ۱ 
© تقدم تخریجہ فی الحدود. 
مم شراب وی یک عداورشر؟ را 


مر ےل یآ کو یں پٹ ہے ےک ہاگ رکو ی مسلمان شراب پا ےو ش لاعت یس اس ا زاکوڑے ہیں »اہ پخ سے اے 
نشہآۓ ادا ےکن شراب اب یک و م ین مدان ےج ےک حد یٹ اک ش سے جو ایک مت 
شراب اس ےکوڑے مارداگر دوپارہ پیا ےا پچ رکوڑے مارو کان اتی ری دق بھی وو شراب پا ہے اور اک برک عارت سے باز 
نو سک نات ا بم ہے ےکراے کر ووی ابراۓ اسلام می جب رکوترا مقر ارد کیا اٹ لوگو ںکواس سے باز رک او رت کی 
ات اور مارت پرا کے لج کے سا تج اس ےک یک یا کیا 2 اور دوم وڈ ے لے عاے کے بع ری باز ہآ ر 
تیر دقو رف یکافرما نبھی جاریی ہوا ھا لین بعد میں اس فر مان می تیر ب یکر ےکی وا نیع مکومفسو کروی گیا اورخود ہی 
اکر ٹیا کی مو جو دگی می نتیمان ن یک کو پا رم تبرکوڑےککواۓ بالا کی وا دیل کر سے جو ائے ےم 
ضوح ہو چا کر 

ایک دور صد مث سآ پک ارشارگہای ے لایحل دم امری مسلم إا باحدی معان ثلاث ن تن 
اسباب کے علادہ چو کی سبب سے سلما نکا خون علا ل ہیں ہے اوران تین اسہاب میں شرب نھ رکا تج کہ یں ہے ای ےکی ۔ 
معلوم ہوم ےک شرب قر کے حل ن لاک شور ہو چا ہے الہتدکوڑے کا ےکا گم بای ہے اورجخرت فاروقی اشم و کے 
زان خلافت یش ال بات پ اجماغ ہو کا ےک اکر شرا فی آزاد ہے تو اسے ۸۰ روڈ ے کے ہا یں کے اور اکر د٤‏ خلام ہو , 
روڈ سے سییر کے چا یں کے اور اک مقدا رکم ن کراب الد ودش ںی بیا نکیا ہے- 
رالتايع أن اليح ج برا وتران لني ين توت رة لافقا بعد ربا ر آله يح في ما لم 


سے وع و ے 


سر مِنه على مَاقَالوٰاء لن الْحَةً بالْقلیْل ليل في التي خَاصَةلِمَا دَكَرنَاهُ وَهٰذًا قد طبع. 


تتجد: ور بت ىہ ےکہ یکنا ھرس میں 77-2 جوم قصمت 7 7ھ 
ود ا ےئ کے کے لی مان پا موک شراب ٹیل اس وت کک میں مارک جا ۓےگیا ج بک کک شرا یکوائس سے نش ہے ء ۔ 


انالا جر اکا بن RA E‏ ہی دای اغیاء کے مان میں 
جیا٣ RE‏ ج ے جح دکا .ھ297 س ان ا ہے جم ا 
کی ہیں اود یش راب تدبا یگئی ہے۔ ۱ 
کی ول ٹر پک م 

نات میں رک ےتا کون پش ےکی سج ےی رکون ا یں 87 
سے اا کم اول تید یکی ںآ یی جس طر متا سے پیک رحرام ہے اک طرں ع کے بح کی ام ہے کین اور پا 
خوت رمت سے مائع ق سپ کن مت کے خابت ہونے کے اح دای کے لے را اور مات منڑیں سے اور ورت ستل ر 
حرمت جو لئ عفر یک اھت کنل وہ رت کا فائکدہ ہہ وگ کہاگ 
کوٹ یف شرا ب معو کو ےگا ل جک وہ نے سے ست ن ہوہوجائۓ ال وق تک اس پر حد پار یں موک کوک رزیل ی 
کیرک ہاب دائی ہونااوشی کا مو جب مد مون شرا باق اور کور کے بے پ نی کر کے ساتھ ای ہے اوشھر چک پک یئی ےہ 
اس لے ا کا شراب ال ےم سےا وت سے سک 


عار جوا تحْليهَ َال جلاف الشافهي ماي وَمنَة سند كر من بعد إِنْ شَا٤ا‏ اء اله تقال هلا هو الکلام 
فی الْکمر۔ 

تر :ادرو یں بک رکوس رکے نان کاجواز ہے اوراس میس امام شی لے پٹ کا اخطلاف سے تج ےکقر یب یم میا نکر ریس کے 

بییسار یشو ترش 

را بے میں تب می لکرن: 


ر کے تلق مرباح شرہ میس سے ہے وسوال او رآ ی بث سے کا عا کی ےس کہ تما سے ہا ق رکا سرک بنانا چا تر 
ےمان امام شاق وڈ لیر کا اختلاف ہے اس مک ےکی وضاحت ای جاب کے اخ ری جیا نکی ہےء لہا آ پتھوڑ ابر ےکا م لیس 
انشاءائشد گر نات کے بح دوہ سب بج ہآ پ کے سان ےآ ےگا نس ےآ پ ی اورشتاقی ہیں۔ 


£ 
ےر لے ہے 2۴ھ *3 


سے سے ےھ المطبوخ اُڈئی طِبْحَة وَیْسَعّی البَاوِق وَالمْتَصّف وَهُوَ 
: بخ فكل ذلك حرام عند اذا غَاَ وش ود بالرّند أو اذا اة عَلى الا ختلاف. 
تم : او راکو کے شیر ہک جب پابا جاۓ یہا ںک کا کادوتھائی ےم بوجاۓے اوراے مول ی جائۓ ے بائ کہا - 


EE DE بت‎ E E E 
کہاگ پیک د ے یاجب تیز ہوجاۓ (امام صا حب اورتخرات صا یں کے )اکتا ف پر۔‎ 


ا نال بر0 ا ا ہے وی اشیاء کے بیان ان 4 


اللغاث: 


اتخلیل) سرک بنانا a‏ إل 0000+( 11 - والباذق) اگورکا 
شر تج کا دای ےک کک ہو اگ جو ارے۔ شعت ف بدہاۓ۔- 


بال اورمنصف فک منص کا م : 


اام تہ وری وی نے ایتدا ےکتاب مم الاشربة المحرمة أربعة کےفر ما نگرائی پار 
یں رار وی ہیں اب یہاں سے ان می سے دمر ماو یا نکر د ہیں ج کا ال سپ ھک اک کور کے شیر اوی ترارش 
پا جا ےکا کے دوتھائی ےکم عق ارم ہوجائے ت یی جس اسے باذقی اور قاری می بادہ کے ہیں +اود اک اتی دک ایا 
پا ےک عص ر کت بکی نصف مق دار تم مو ہا ےو ا ے منصصف EE E‏ 
ناما اعم یی کے بییہاں جب ان میس ج یراک س یہ ہمد ہس ہت 
ھجت وت : 6 


تووس۔ ی وھ کت رف و تا 
وَقَال راع ا انه ماح وَھُو قول عض المعتزلّة أنه مَشروْب عيب ولس بحمرء و ا ن رقیق ما 


و ےر ەرو رعو ي ردو د 


مطرب َلهٰدا بجتمع عَلي الفاق فیحرم ‏ مر فقسا الق به. 

:ام دد الف رات ہکا ہے اویل کیال ےا ےک شرب چ ر 
۱ نیس ےء ہماری یل ی ےک بے گی مو سے اورلزت داراورکی فآ گی مول ہے ای لیے اس ضاق جمس درتاے:(زا 
اس تلتق جا تا 


الات : : 
۰ ڑھباح ب4 جال طالءعد م١‏ اھر 0 ۷,۷80 ۔ ملد لزت شرحت 
وسرورانگی_ ظالفساق کچ لیے 


امام اوزاگی اور شرع یکا اخ ف: ہ8 
فرماتے ہی ںکہ ہمارے یہاں ظ با ذقی اورمنص کا پیا ام ےکن امام اوز اک اور بشرم لی می ان کے پیٹ ےکوعطال - 
اورمہا گر وا سے ہیں اور ول بی لک ہے ہیں کی رام ہے اود دوفو رکش ہیں ؛ کک ایز شروب ہیں ای لیے ا ن کا پا 
۶اک و جار مل بی ےک شرو بکمو گاڑھا سے ج بک ردوفدں رق مون ہیں ان مم لزت ہو اوران کے 
چ سے انسان د موی طا رک ہو انی ہے اوردہکیف وسرو کے مام مس جا تا ہے ای ےم د ھت ہی ںکرا نا پنے کے لے 
فمائی لا کے ہے ہیں اورا نکی دکاوں پر ٹیا دک مما ر تا ےہا ان ےکی فیا تاق سے اور ا یکا ازال راک وک ہکا 
جب شی تام قراردید یا جائے اپ ادج فساد کے تش نظ ریہ دونو ں قرام مو گی ۔ 


7 ۱ 
و نای © تو ھا ایک پٹ ال اشیاءکے بنا 
۔ کی کرد رزظ۔ر الاو رو دو و ى ہور رر رڈووق ے سے و۶2 وو 
وما انيع التمر وَھُوَ اسر و هو الئيءُ من مَاءِ التمر اي الرٌطبِ هو حرام مرو رال شَرِيْكَ بن 
سیر رٹ گرا ور حت ن ع ب وخر الحرم تخل ر 


2 اد ووبلا yT‏ 


اِجُمَاغ الصْحَايَة ینان غل اا رالايّة محمولة على الابتداء وكات الاشربة 


او و مورد 


مَاحَة لاء وَقِْل اراد به العو بح مَعْناه الله اعم دون من سرا وَتَدْعُوَْ ررق عَسًَ. 

١‏ تتجد: : ری یق تاور و کر ے ج کدرا ورو ں کی انی ہوتا ےو بیترام اورگروہ ےرک ب نکد اٹہ فر مات مہ کہ وہ 
اع ہے اس سے ےک اشر تیا یکا ار وکرائی تم لگ اس سےکراودرذق سن ہناتے بوال تھا نے ا کے ذ وی دم راان 
ایا ۓۂ عالاکگ ہکرام یز سے احمان جت شن یں ہوتاء ہمارکی ول حقرات صحاکرا کا امام سے اود اس بر وو حدی کی 
ولال کر ری ہے ے ۴م اس سے پیل رای کر چیہ ہیں ء اوآ تکر یی ابتڈاسے اعلام پول ہے اور اس وقت تھا م شرائیں 
م تیاو ی ل یسپ کہا ےق اد اود کامطلب بی کرت وگ ای ےرا وار اروز 
دة ہو۔ والل ایم 

اللغاث: ۱ 
قي پ اف مہ لکشب وع پاٹ .حر 4ازکا۔ 


ای عبارت سے شرا بک تیر ی مکا ان سے میں کا اگل کل" آدھ ورو ںکوزیادہ دن تک 0 
مس چاو ےر سے سے جو جو اورر نک اور ما ےا ےش تم کون مات یہاں ا کا بین ام اور 7 ٹین شر 5 
ین عبداوشد ویره کے بیہا اش ت رعطال اور صاع ہے ا نکی دی لق رآ نک فان ے وتتخذون منه سکرا رزقا حسنا ے 
اںآیت سے ال کا است رلا ل ا ی طرب ہ ےک ال تتا نے ال سے پل ومن ثمرات النخیل والأعناب را اے اورتھرات 
ل اا ق ال جا ےکی راقع ووی علا ل اور مہا موی ؛ نچ راف تیال نے ا ںآ ہت 
کر یہ بی ای تو ںاوخ رک کے بنروں پر احمان جنلایا جح مت سے احا نکیل جلا ے ءاپزا 
ا جوانے ےکی تی قری عل وت مر لے 

ولنا الخ فرماتے یں کش ا ریا کاک امام ہا ری رل ہے یمن عبدارزاق ین کاب 
د یکو پیٹ یش درد ہوا اورطیب نے اس کے لیے سک رکھا نا جو کیا اس بر حرف عبدالل بن عو نے فربایا ان الله لم یجعل 
شفائکم فیما حرم:علیکم نی بس چکو او ن ےت برا مکیا ہے اس ٹیل تھہارے لیے شفا ھی یں ری سے اس سے معلوم ہوا 
ک کرام ہے او ررر ے نمی ے اپ زان 2 حر بھی حرام گی اس کےعلادہ الخمر من ہاتین الشجرتین کے الفحاظ سے ال 
سے لے ج وتم میٹ ث یا نکر کے یں دیع ترکی رمت ولال تل سے کوک الشجرتين ES‏ کے درشوں 


ہے بر پر مر AL‏ تیر ii‏ اشیا کے مان یس چا ۱ 
کی طرف اشا کیاکی تی ہاش تر را چرنہ ہوک نق رک طرئح ضرور موی او رق رتام ہے اپفرا کک اس کے قرجب قرب مول » 
ای لیے عبارت میں رام کے بح وکرو ہکا اضا کر دیا گیا ک علوم ہوجا ےکی تھ کی م خر ےکم ہے۔ 

والآیة الخ صاحب برای شیک ین بدا کی جن کرد ہآ تک یہ تتخخذون منہ ال خکا جو اب دےے ہو فرماتے ہیں 
وک ای رط رک اباحت بے ات دلا ل کنا درس ت نیل ہے ءکیوکمہ ےآ یت ایتا سے اسلا مکی ہے ادر اتر سے اسلام 2 می ات تر 
کیا خوش رھ صلا لی فرور وو بعر میں 2009 ہیس اس لیے ا ایت ےآ کر ا 
ب 

نف لوگوں نے ا ںکاایک جواب کی دیا س ےک آ یہ یکر یہ یٹس فو اور شقاء خد او رک ےس ےک ا ے لوگو اٹ نہیں 
انگوراور گر کےپپلوں سےنوازا ےا نتر لیک چاتطر سی سے ا کا استعا لک نے 003 بتوں ے استعال 
کرت ہواوررز سو نکچ و زک را ع نا ہے ہو۔ : 


لئے 4 رز 1 کے 


وے ۵ اٹہ 
راما يع الربيب وهو الي ءَمن قاع الرّبیْبٍ فهو حرام رکا شڈ قاد رتاه علث ارتا اش 
کڈ گا لی بن کہ ر9 أن رنه هزو اذ شريَةه دون تة ار حتی بِفر تجلا و د 


و9 او پور مس وے اود 


تل لان حرمتها اد حرم سرت سے ختی یسگر و وجب 
بشرب 7 الکمرء وَنَجاستھا حَفيفة ة فی رواية وغَليطه في أخرى وَتَجَاسَة الحم عَليطة رواية وَاحِدة 
ر چه: اور ری لقع زییب ششک ا ف ہاو جب وہ جیز م وکر جو مار نے کے نو رام سے اوراں می امام اوزائی 
کاانتلاف اور ول ای سے پیل ہم یا نکر گے ہیں کان ور ےتک ہے یپا ت کک رای علال 
نے وا یرسکی جا گی ج کن ماوعلا لکن وان ےکک ری چا ےگ اوراس لی کان شرالو کی حم ت اتاد 
ہے اور رکی می ےے اوران کے ےج ون واجب موی یہا لک کہ پٹنے دا اونش ہو ہاے اور شرا ب کا ایک فظرہ 
بے ے عد داچپ ہل اور ان شراہوں کی خجاست ایک روات کے مطا تی ہا ست خخیفہ سے اور د وسر روابیت کے مطا ٢ن‏ ناس ۱ 
فا ے جب کا یسا 


اللَاتٌ: 


پڈالنیی یا طاضتة با مخت ہدنا۔ خلا یہ جو مارناءابلنا کت سے 
کی ادرک تیاس ۔ وا خلیظ تاور زا وش ھاس 
پش یشرب تم الزبییب اوراس کا ۲ 

اش بجر اقام ادل سے ی چت ہج کا حامل یسپ کش ارم کا کیا پا رج ہو جائے اورا ٹیل 
جو لآ جائے تذ ہوارنے یہاں ال کا یا رام اور ائ ےلکن امام اوزائی ٹڈ کے یہاں اکا پا درست اورمباع سے خرن 


A rt AFR DIOR De iy 
کے ولاک وو ٹل ھل مآ کے ہیں اس لیے بیہاں ان کے اماد ےکی چنداں ضردر تی ہےہ ہاں ھال ہے بات ذ کن یں‎ 
ر ےکر کے علادہ ازن منص ف بقع تر اور ڈیب دی ہک توم ری رمت س ےک او موی چ اور رادرک اشرب لا‎ 
یش جاردوج ےر ے۔‎ 

(۱) خمرکیعلا لکن والاکافر ےکن در اش راوطا لک ردان والا فیس ہے۔ 

(r)‏ رم یپ ے دش یہ کاو تاب دنت ام شا ےب بچ جک رش کی 
رم ی اوراماری ٤ے‏ 

(۳( رارق نکر متا ری اگل سے ی س ودک مان کرو کے پیا ے 
ای دنت مد ہار ہوگی جب ہے دا اوت شآ جاے چنا ما ار یی والےکونشینی ںآ یا تو اس پرعد ہار یاس ہوگی۔ 

)١(‏ تافر ق یر ےک نرک ھاس ت ھاس لت ہے ال س کی ک افا فک ہے اورصرف ایک بی روایت سے جب 
کہ ویک رشرابو ں کی تھا ست سے تخت دو روایتیں ہیں :الا ایی میس امیس ناسر غل کہا گیا ہے اور دوسرکی روابیت یس ا نکی 
ناس تآونچاست خفیف کہا گیا ے لیا جب شم اور وکر شراہوں یں ای فرفر کر ہے نے فلا ہر ےکن کی حرمت ان شراب ں کی 
ی ی اون کے کان اون کی نے کی ور ول 


تر رر رج ا ص سک کے ¢ وہ ج0 سے سے ا 2 ر 
رجور بيغا يضمن متلفها عند بي خَبقَة نأ ا لما فِيْهِمَاء اه َال متقوم وَمَاشَهِدٹ دة 
1 یا ولو ر کے 9 


قطمية ب بسقوط تقَوّمهاء بیعلافِ الْحَمْر يرأ عند جب يمتها لامها على ما عرفء ولاینتقع به 
7ی بب و بب 00 هب بالطیخ أَكفر مِنَ 


وور و 


الیصف دون التي 


زچه: ذ اورامام ااولیفہ لچ وٹ ھی کے بیہاں دگر اشر کی ق جات ہے ادراکیں ہلاگ کر نے والا ضا ہہوگاء؛معخرات صا یں میب 
کا اورضان دونوں میس اختلاف ہے (امام صاحب 2 ھی کی وکل ہے سے ) اس لی ےک ىہ مال توم ہےاوران کےتقوم کے قوط 
پو ی دنل اہ ہےء رضلا فر ے۲ ہم امام صاحب وی کے ہاں ( حلت بے )ا نکی EET‏ 
یی اک معلوم ہو ی اوران اشر ےکی کی ط ر کاکوئ یٹفیس ص کیا جا ےگا ال ب ہک بیقرام ہیں اہم ابو لوست رر 
ہے مروگ س ےک اگمہ پکانے نتم ہونے وای مق دا رنصف سے زیادہاور لٹ ےم ہوقو ا نکی کے چا سے۔ ۱ 


تر کےعلادہ دی رین شرابو ں کی ع ویر ہک اوراخلاف: 


صاصب پ ہرایہ نے اس عبارت می قراو ر وکر اش ریہ کے درمیان ایگ اورفرق یا نکیا سے اواد یے ےک متفقطور بر سب کے 
یہاں ترک ع پال ہے ج بک امام ام لیڈ کے یہاں دکراشر یک ہنا بھی چان سے اور کرک وی یں بلاک ضا کرو ےا س 
سے مان لین بھی جات ےش اس رصان واجب موگاء ال کے برغلا ف حرا صا ین کے یہاں دان اشک خر ید وفروشت . 


9 ہے E‏ تی کر پٹ لاش ما شی ج 


e‏ پیا ال قوم مین 
اورتی کی در سے می ان سے استتنادہ درست ا آخرا نکی ت کس لیے جات موی٢‏ چا رڈا لے کے لے؟ 
ا م ول کی وسل سے ہ ہک رای مال قوم ہیں اوس بھی وکل سے انا قوم ہوم اق یں ے اپا جب 
ان میقم موجود گرا نکی تھی چا گی اورا نک لاک نے سے لا کی داجب ہدگا ال کے ظا فر ہا ال ١‏ 
) ارم پل اق ماق چا یاک کیبل ے۔ 
غیر ان الخ اک مکل ےسک چب ااا اعم ی کے یہار کے علادہ وکر اشر E‏ ۰ 
یکنا ن طر واجب ہوک ضا ن ی با مان لق فر ہے می ںکہان کا ان مان ق ہوک تما نشل یں ہوک ہکیونکمسلران کے 
لے مال حرام می تر فک رن طا ل کال ہے اس سےا نکا مان لی تمت داجب ہوک ہک ہسلم کے لیے تصر ناش ر ے۔ 
ولاينتفع الخ فرہاتے ہی ںکران شرایوں ےس بھی طرئ کو یع اا مدان کے لیے ہا یں ہے ؛کیوککہ رسب 
عم ہیں اود اہر ےکٹشرمات سے حاص٥‏ لکرنا پا یں ہے۔ ۱ 
۱ وعن ابی یوسف الخ اام لویوت ٹڈ ے ایک ردایت قول ےک راگ را 0 
ے ال کا نمف حرم ہو جائے اا ااك ر موت ا نکی جا تڑے ہکن اما مکرنی ول فر سے می کد روات امام 
دلیف وٹ سے شبورکیس ہے مور دی ہے ج پیل یا نکی چن ئ کاعدم جوا ہے۔ (ہنایا/۷٣ع)‏ 


یا .ت 


توود 


7 في الجاع الصغير وم ذلك هن الأشربة 27 په» ال .هذا الْجَوَابُٔ ي العموم 
الان لاجد في عيرم وھ نل على 3 مَابتَعد من الحنكة ey‏ َالْعَسَلِ را خلال عنة 
ابی ية ايء ء ولايْحدٌ سارب عند ران سکر هن راقع طلاق السُکران من بمنزلة الم وم 
حب عله بانچ ون الما تال ون مکو وا ا را وعد کارا ردا کر م رمق عة 
شکر من كما في سَائر الأشربة المُحَرَمَةٍ. ٰ 

تزجه: اا گر و اش نی نے جا مر میں فر مایا کہ ان چاریں کے علادہ جوشرایں ہیں ان می کوئی تر ج نیس ےب ححقرات : 
ما رما سے می کا موم اور بیان کے ساتھ جائ یر کے ملاو س کک اود کم ا بات کاصراحت ہ ےک ہکہوں: 
ج تشہد اور جوار سے جوشراب با جال سے وہ امام ابوعنیفہ وی بھی کے یہاں طال سے اود امام صاحب ویز کے فان اشن بج نے 
ال پر حدکیس لگائی جال ےگ اکر چہا سے اس شراب ے اش آ EL‏ تر کی ا سی OBE‏ 
یس ےسیا ا وا دی اور ووش جس کیل یک او زو ڑ ی کے دودح سے زال موی ہو امھ ایی سے قول تل امم ےاور 
اہ اسے پیے دالا لے شآ ہے و اس بے ص ال جا ےگی اورنشآ جانے کے بعد ا تو یکی طلا بھی وا ب کے 
ا کک 


مج اکا جلر() FIER‏ ایا یا کر ہے وای اشیاء کے بیان شش ٤‏ 


اللغات: 


طلا بأس بكو 7ں یں چا ہے۔ ا وضاحت راخت 237 بات۔ وإحنطة 4 گرم 
[إشعير 4 جو [إعسل پشہد الذرة ی البح ہہ بک الین الماك وڈ یکا دودٹ۔ 
عارڈرالوں ےلاو درش رالو ںک 
صاحب ہداہہ یا ئح سن رک ایک عبارت میا نک سے ہو ئے فرماتتے ہی ںکدامام مج نچ ھی نے ابی ا کناب میس بی مل ہیان 
کیا ےک باق تراورخیژتم کے علا دشرا بکی اوی اقسام ہیں دو سب علال ہیں اورا یں ہے می کوئی مر نیس ے 
لن بانع صن رکے شار نے ںک اشر ہا اہ کے علادہ ویر شرا ںان تک رضخ کے اھ ہا ع ضف ےار 
نہیں او رعلا لن کیا یا سے ادرا مک وٹ نے جائ نم چوک ام نشم وی کی مروبا تکوش کیا ہے ہجام نی ری 
صراحتہ ا با تکی وضاح تکر لی ےک امام م شیا کے یہاں اشرہہ ارہ کے علاو ہگیہوں جوہ جوا اورشجہد وغیرہ سے با 
جانے دای شای علال اور میا الاستتھال ہیں اور اگ رکوئی مسلمان ان جس ےی کی بی مون شراب چچتا ےا اس پر ھکس 
اکا جا ےگی یز اگ کو یندم ویر کی شراب ف کر لے مست ہوا تا ہے او کرای عالت می ابی یو کو طلاقی دبا ےت 
ا یکی دک مو طلان داش نہیں ہوگی اورجٹس طرں سو سے مو ے آو یک طلا س وال موی اور بک پا و ڑ ی کے دودے سے 
نے میں مست ہوجانے وا ےو یکی طلاقیننیں وا موی ای ط رح اتکی طلاقیبھیننیں وا موک صاحب محیط نے بھی اس 
و لی سی ے۔(یلے) 
وعن محمد ولف الخ فرباتے ہی ںکرشرا بکترم ویر ک تق اہ و کا ری یہ ےکن کی طرح دی رام 
ہے اود گر اسے پیٹے وانے بنش طارک ہو چائے و اس بعد ہارک موی او راہ ای نش کی حالت یش دوطلاق د یر ےآ برا کی طلاقی 
بھی وا موک :کو کہ اما مھ ول ندم ویر ہک شرا بکڑھررقیا سکیا ہے اور ای کے لیک یکندم ویر ہکم اہ کیا ہے۔ 


“Af‏ 7 اھ ہج 7 وب ھ2 a‏ ص 
e‏ > الث باب 29 : َ ولایفسد فان 
ٌ 7 وو و 3 


اڈ بل ریہ تو شی کال بل بن ذا کت 
9 کب 0۳۳۷ھ" 
الله ء عا وار ا ية الو علی الح اَي وره فيما يحرم أصل شربه وَفِيْمَا 


ر3 و لاو ردظطد و ےر 9 


او ا ۱ 
e‏ تقال واس ڈب ۳ حیبق راید 


ّم حرم کل مُسکر وَرَجَع عَنْ هذا الشرط أيضا 


ج آفابل عیککمواص E‏ رید عسیر 
رجه : اورامامحھر واو نے ہا صن ریس کی قر ایا ےک امام لوست لیڈ یف رماتے ہی ںکہ جمشرا ب ج مارنے ھر 
ری دو ں تک إن ر سے اورت راب شہ ہو یل اس ےکر و متا ہوں پچ راکھموں م م وای تول طرف رج کر اکان 
ک پہلاقول ما وی سےقو لک طر ب ےک ہرنقہآورترام ےکر ابا مالو لوست وا اس را مل ترد ہیں اور مامح ول کے 
تول بلغ 6ػ ے یغلی ویشتد ( چو مارے تز ہوجاۓ )اوران کے تول ولایفسد کے یں رلایخمض 5 
اورا کی وو کے اخ راس رت کک شرا کال ہا ای کوت دشر تک زین ےڑا بی اس ےترام ہونے 
.0۰ سےا یط رر روک ے۔ 
اورم اوی ول ای مدب قیقی شد کا انت رک سے ہیں ےم نے اسک یش بیا یکرو ہے می نا اصع شرت 
7ا اور کاک رام ہے اوراے م بعد ںی انشاء اتال پان کر یں کےءاورامام ابولیسف وا نے امام الوضیفہ ہی 
قو لک طرف رجوںغ اپا رن نے ب کو یں تر اردیااورا ی شرط ےکی رق اکریا۔ 
اللَات: 
اشرب شر بک تی ی شرب برو تج بی جاے۔ ردپ مد وناے کنا تر ہا ئ مض ہہ 

کیٹا ونا مرش ہونا۔ ۱ 


نام ابوبییٹف رٹل ک ای ول اورا 91 ےرچ 
سور تہ ےکا سے ہا ار اناگ یکا کب "9 0 


ا ہیں جو اور تھ زی کے بعد دں دفو ں کک باق ر ہیں اوران مم شکھطا بن یا او کو غر ایی ہآ کے تو ہکرام ہیں ء پک رنھوں 
نے اپنے اس قول سے ابام اشم ول کے تو لکی طرف رجو عکرلی اود اک بات کے قائل ہوم ےککہکندم ویر ہک شراب مرا میس 
ا ا ایک تول اما مھ ولچ کے تو لکی ط رح ےک ہہ سحقرام ہے نی ان کے اقول کے مطا بی ہے 
ر یں ترام یں کرای شرط کے اتک جب چون اورشرت کے بعد دی دنو ںک تک اک یں یکن امام مجر ویز کے یہاں لے 
راش ں حرام یں پزا اگ چرام بو بیس ف کا قول ابا مر میور کے تو لکی رح تھا یکن اما مجر ولیہ کے مہا کشر ایا مکی شر یں 
یئ رای ے ”ال آنہ تفرد بھذا الشر ط“ یں ہام ابو مف :لیے ال شرط س نر اور وحیر یں ۔ ) 

ومعنی قوله يبلغ الخ فیا ہی کہا مابوییمف بل کا تول يبلغ یغلی اور یشتد کے ٹل ےاور لایفسد ۔ 
کت ےی بس ہے اور ظا ہر کہ جب شراب جو اورت زی کے بعددل دن تک با رےگی اورا شی کاپ نی 

آ ے٤‏ ۶ یقن نی ادرزیادونش وروی اوسر ہونا ہی اس کےترام ہون ےکی کا 

ومغل ذلك الخ ن امام ال ولوف بی کے تول کی طر یی ریس افر بن سینا این عا سے مرو ہے اور ان کے 
کلام ٹس اس بات کی طرف اشمادہ ‏ ےک دس دو نک ککی بقا +شرط ے۔ 

وأبوحنيفة الخ ا کا اکل بی ےک امام انم وھ راو ریز وگ ٹس اکل شرت اور یقت شر یک اتپا رہ ے ہیں 

- مین ہو ا نیز ارا می شرت جوش او رچ ھاگ پیا ہو جاۓے و وہ ترام موی ور شال لپا برا ےکی ارت علی الحد ے 


ہے دای اشیاء کے بیان میں 


RA وی‎ I 
ے اک طرں فیما یحرم السکر منہ ےق آوزشیز‎ e شرت اور جو ویره مراد ے اور فیما يحرم أصل شربه‎ 
در مرادہیں-_‎ 

وابویوسف تاغل الخ فرماتے ہی ںک امام اورسف بنا لے یی کے تو کی طرف رجو ںحکرلیاے می زش رہ 
ایام کک با رت ےکا شرط ےکی حک ریا 9۰ تھی 0۹۷۹8 
ایام کک بقا شرط ے۔ 
ر بي ل صر وَلِيْڈ مر وَالِیْبِ إا طبخ کل راجا مهما ئی بحو حال وا ا لذا شرب 
من ميلب على یہ آنه ليکر من عبر لَھُو وَلاطربء وَھھٰا ء ہت 

ايه مل حو بای رفوي مااي حرام وگو کلام في امل التي نره 

شَاء الله الى . 
زچه: اور ابام تہ ورک ویو ےکر الق ورک میس پیش یا ےکر و ای کاک موی ن پیا گی تو علال 
ےا اکر چ جو مارے بشرطیکہ اس میں سے ات قدا سپ کہ ای ےن بر الب ہوک یہو وسرور کے پیر س7س 
را تین بے کے یہاں سے اور ابا مھ وای وشا ق ول کے بیہاں ترام ے اور ای یل وی بث ہے جو شای بس سے 
اور حم اسے انشا ءاب تیال ییا نکر ی گے۔ 


2 ار 


ورت سنلیب ہ ےک امام فد ورگ وم ےس مد 
والا اس مقار یل ات ہے ےک بو وسردر کے غ راس کے نے سے نش دآ ےل حرا ت ین با کے یہاں ا کا یا علا ہے 
رويز یز یکیوں نہ ہو جائے ان رات کے یہاں ا کا پیا علال سے ج بک اما مہ اتو اورشا ی ون کے بیہاں ےکور ہ 
یکا پیناترام ہے دراصل ب اختلاف اور ای کے مہا حث اس امطا فک ایر ہیں جوحعی اکور کے انے کے تلق سے جب ایک 
دومث تم ہوجاۓ او تم ا ےآ کے چ لک ہیا نکر یں گے ۔ انٹاء اش تھا لی 
ا ٹم وسو ا 0 72 کے ہے 7 کر ٤ہ‏ 5 وت 3 ي 
قال وَلاباسَ بالځَليطين لِمَا روي عَنِ ابن زيا انه قال سَقَاني بن عُمَر د راكذت اهدي إلى 
ُمْلي, فَعدَزْتٌ اله مى المد قأخبرتة بذك فال ادناك على عَجَوَقِ رت وَھذا مِنَ الَْلِیْيٍْ وان 


روو 


تح ن اوي عله مرکم ارب وهو ايء اوي ائه © عَليْه السام ر لی عَنِ الَْمُع 
ين التمر وَالَبیْب والرطب وَلیُسْر مَحْمُوّل على حَالّة اة ركان ذلك في الإبدآء. 
تر رتےے۔۔ ےت ےڈ 


7 نا صلی جلر(م) AREA EHD‏ پینے وای اشیاء کے بیان شش 5 
نے الییاشریت پلا کہ یش ات گم کے ےب دی تھا ؛ چنا را گے دن مج ان کے پا گیا اور اس وات ہکی اہی ں خر وی۲ 
ھوں نے الاک سے تھے داو شس پر اضافییی کیا اور یخلیا 20ئ0 اگ اس س ےکحفرت ای تر سے 
ور ا و کر رف ر اور 
کور ی وراو کدرا چو رکو کر نے سے لے فر مایا وہ تیا یکی عاات کول نے ای 
للَات: 
تمر ےجو خر ہیبش نیز جور اش کا پانی۔ ولھ پیل تاشا۔ بط رب عیاش ء خی 
#الغلت ابی )اورک شرا ب سک دو ٹم ہوجاۓے۔ 
تخرنج: 
0 اخرجہ مسلم فی کتاب الاشربۃ باب کراھۃ انتباذ التمر» حدیث رقم: ۱۸ء ۱۹. 
کو راو شش سنوی مرو کا ٠‏ [ 
ابی مت تلو یا ےق لای اورک سکی ہو جیورت ستل ہے س ےک اک رکو ف چو راو رش کو کر انت اورت ملا 
کہ اسے باکر شر مت پیا ےآ یہ درست چا تز اور لال ہے کیوکہ این زیاد سے مروگ س ےکہ یک مر حفرت اہ عم رجا نے 
ھی ںبچوروو کشم ش اکس جو پلا یا تدا نکی قل تل ہوئی اوران کے لے اس ےگ ہا مکل ری ؛ کو کر اتھوں نحطت 
ان عم رٹ سے بے داقہ نا ھوں نے فربا کہم نے ت صرف اد کھو راو شش اجس شر ہت پا تھا جو چا ہوا ھا ا داقو 
ےمعلوم ہوا اکر سکرنے کے بعد چا بھی لیا ھی اسے چ کوٹ مر نی ہے ور صرت ریہ کی آدی بر گے 
کا م نہک رتاء اس لی کم خود ان سے ےش کا کیا اور ایر ب ہوا پا پلا سے اور یکی مت مردئی ہے لبا ا کا چا ہواغلیا پاات ای 
کے جوازکی وکل ے۔ 5 
وماروی الخ ا لکا ماگل ے س ےک ایک عد یٹ مس جو پان ےت راورز یب نی زگمددائی اور کی ہو یمچجورو ں لوی 
. نے سے فر مایا سے وم نعت وای تھی با عاشچ تھی اورقیا سا لی کے کیش ری او مہات کا مقصید ےت کے 
ایک بی طن 170ئ0 بت بن اکپ تاک دو کے غر با کی اعا مت اورت رت ہو کے ؛کیونکہ ابر اۓ اسسلام میں لوگوں 
الاک اعت و ن کے رورت مور جھے۔ 


وی و ی و و 1 

قال ويد لعل وَالتيْن ويد الجن وَالذرَة وَالشَمِیْرِ لال وَإِن لَم یم » وهلا عن أب عَبْقة واي 
واي يوست تم اید ادا گان مِنْ َير له ررب قز © عَليه السلا م اْحَمْر من هَاتين الشجرتين وسار 
الى الكرمة والتَخلّة» حص الحرم بها وَالْمُرَاد بيان الحم . 


برتجد: فرماتے ہہ ںک ہد اور اک رکی یز او رگہولء جوار اور چوک نیز علال ارچ ا جاے اور کم حرا ت ”رن 


ج ناب تس یکس7 روس و بججوری .دص“ عممرر 
ا کے یہاں سے ج بک اہو ورور کے ای ر ہو اس ل ےک ہآ کل کا ارش اکر ای ہے نھ ران دودر خضل ےن ہے اورآپ نے 
اگوراو مور کے ورشتوں کی طرف اار:فر مایا وگو کے پٹ ےترم :پک ا ر اا 2 اك 
کرناے۔ 
اللغاث: 

لبيد امسلپ دک و لسرم Ck‏ ۔ [الشعیر چ جھ۔ بکرم چ ائو رکی تال 
لا نخلہ ورگا درخ _ 
0 تقدم تخریجہ تحت حدیث رقم (۷). 
لف نیزو ںکا اورعلت: 

صو رریی ستل یہ ےک ارو ت ہر اورا رکا رط پنیا ے اندم جاور جوا رگاس شربت پیا سے مرا ات ین 
ا کے یہاں ہہ چا تہ اورعطال ہے اور اسے ہے می سکوگی قاحت با اا اہ چ پاۓ !خر پء الہتہ اتارسیان رے 
کیہ یڑاہو وسرو سے عارک ہواورقوت پر اور اصلاح مکی غیت ے ایا E EE‏ 01 کات 
”الخمر من هاتين الشجرتین“ ادر ای عد یہت سے وج اتد لال ال طور بر ےکآ بل اکور او رور کے درضتوں کے سا تھ 
تب مکو ان فر مادا ے لپا اگ اور اور کے سا وی چ رکو اکراورخبطا بن اکر پیا جا ےگا تو اس ےرم تخا ہوگی اورصورت 
سیل یں چوک پر اورا یر انرم اور جو ویر ولا نے اورک سکر ےک ستل ےہ اس لیے اس سورت بیس مرکوروشرااوں ےر مت 
ان یں ہوکی اورا پیا درست او رعلا ل موگا_ 


م قل یُشَْرَط لبخ لاناحیہ وَقيل يشرط َھُو الْمَکُوْرْ في الاب ن ليه لدعو إلى کیبرہ 
كَیْفَ ماکان . 

رز چه: یر ایی قول ہے ےک کل وغیرہ کے فلی رک اباحت کے لے اسے پاتا حرط سے اور دوسراقول ہے ےکہ پاتا شرط 
یں ہاور یناب میس کور ہے اس ل ےک اکال اس ک ےک رکا ای یں مو خوا دی جوا گی۔ 

تقنحخ: 


نت کا ا ان کش رط ہونے امہ ہو نے ہللا 

0 ہلاو ل ی ےک ہمت شرط ے اور بدون رخ کور خلیط علا لش موی _ 

0 ا ویستي سان تن ر شر ہیں E‏ کے خی بھی لیا اوریڑ علال اور چا ےء 
ییک ور م بھی ہے اورا کی وکال ےکھد ومر ہک خی لی کی طرف دای کاں ہوتا خرادوہ کی یا کی ت مدای 


الال جلر(ع) SERA J‏ ہے والی اشیاء کے بیان ں 8 


لیےاباحت اورعدم اباحت شں وی ےلو فر کس ہوگا۔ 
وهل يُحَذٌ في الْمْتَعَذْ مِنَ الْحبوّب ادا سكر من قل ليخد وقد د كرتا الٰوَجْة من قبْلء ا 


2 ا م ہے سے ہے 4 و ہو ے‎ eb, 

بح ل روي ن کر اااي ينن سر ون الذْرن ته يد من عير فصل > وَهٰذَا لن الفسّاق 

َجْتَمعُوْنَ عليه في رَمَاننَا ِجْيمَاعَهُمْ على سائر ال ية بل قوْق ذلك وگذلك المد بِنَ الان اذا 
a>‏ بے دم ہے وہہ دہ یہ ثے> 2ے وج اه درت ےد وہ 

شع هر على هذا ويلإ المع بن لين الد ك لاحل عند ابي حنیفة ِا اغتبارا بلحمه اذ هو 

2 لو ےےل کر وا ا 

مود ِنهہ قالوا راصح انه جل لان كرَامَة ر ٣‏ 

ود تی إلى لہ . 


رچه: : اورک گیہوں ویرہ سے بناگی موی شرا اب ہے دالےکوعد ارک جا گی جج بک را یکواں سے نش ہآ جافے؟ ایک قول 
کےا ےھ ن ی ا کاو ی رسکی کل انکر کے ین کوت ع را رن ےب 
۱ ای جا ےکی چاچ تھ لی سے اش کے مق مدکی ہے جوشروں سے نٹ ھآ جا ےکاسے عد ارک جا ےگی کی 
تخل کے اور ہا دج سے س ےک مما ے مانے نل فاق اس برع ہے ہیں جیسے وہ دن رشراہوں ی مو کے ہیں براسں سے 
بھی بڑھ چٹ کر ہاں کے کل ` 
۲ اورا ہے ہی دودعمول سے بنائی جانے والی شراب جوتیز ہوجائے تو ووی سی عم پر سے اورک نیا ہکھوڑ ین 
نای جانے دای شراب امام اب وعفیضہ ول کے بیہاں علا کیل ہے اس کےگوشت ب تیا کر تے مو سے کوک دود مگوشت بی سے 

پدا ہوا ہے لیکن مشا فرماتے ہی کہا کک ےس کہ دشرا ب کی لال س کیرک اس کوش تک یکراہت اس لے ےکا سے 
با قرار دہ می شال“ چھادکیشخمکرنالاز مآ ہے ی( گوش تک یکرامہت ) اس کے اتترا مکی وچ سے ہے اپا ای کے دود کی 
رف تعر ی ہیں موی _ ٰ٘ 

پا متخ ےچ نایا ہواء اکل کیا ہواءکشیدکیا ہوا۔ و الحبو ب یہ دانے ءاناغخ ءفلہ- 
ندم جو وتر ہک شراب کےنشہ ب عد مگ کی اکس ؟ 

عبارت شل وجوب عد کے جوانے سے دومکے بیان کے کے ہیں۔ 

0 کروی گرم ج اور جوار وٹی و کی بی موی شراب فی لے اور موی ہہوجاۓ فے اس پر صد جار موی یں ؟ 
فرماتے ہی ںکراس لے می وقول ہیں۔ ۱ 

با تابر وا فر ہے ہی ںکشرا بکندم وغیرہ سے نٹ مس آنے دا ےش وم کیرک س کاضتل 


7 


حم لِمَا في اَاحَیہ مِنْ قطع ماده الجهاد اولاخترامہ 


و لے (UL ORL EYO Ce‏ 
کی کی ہاب دا یں ہوتا اورٹس ط رح بھنک وخی ر ہکھ اکر مد ہو ہونے وانے پر عد پار یی ہولی ای طرع اس کی ع رک 
ج یا ك یں وگ صا تاب نے وقدذ کرنا الوجه سےا ی طرف اخار مگیاے۔ 

O‏ دو سرا قول جوا ج ادر عاس امشار کا اتا کیا ہوا ے وہ ی س کا ندم ون رہکی شراب ہے دالو شآ جا ےو 
سے عد مارک جا ۓگ ء چنا نچ اما مم ای سے مردئی ‏ ےک جس آد کوجھی شراب ےن ہآ جائے اسے عد ارک ہا ۓےگی؛ چنا 
اما سح وت ای سے مر وی ےکچ سآ د یکوک ی شراب ےن شآ جا اسے عد مارگ جات گی خواد اس نے شراب الورک پیا ہو یا شراب 
انی اور ری اف یتقعیل کلعسای وت اروف لا س بی س کہ ہار ےر مانے ہیں (صاح پاپ 
کے مانے میں ) فا و فیارششراب کے پا لھا ی شرا گنی کے زیادہ عاو ہیں اورا ی شرا بک یکشرزت یا ہولت یا پچ راس کے 
مباع ہو ےکی عقیرت کے یش مرا نکی وی اس می پھھزیادہ ہے اس لیے دن فاد کے واس سے نش ہآ نے پر ان شرایوں 
کے سے والوں کی صد جار یکا جات گیا۔ 

© وكذلك المتخذ الخ ایک ای ہے س ےک اکر وووعو نآو بلاک شراب اور لک یک ال جاے اور وہ ای تيز 
ہوجا ےکاے پخ سے اش ہآ جا ے کیا نے وانے بعد ہاری ہوگ؟ مر مات ہی ں کا لے مم سبھی دوقول میں )١(‏ مد واجب . 
وک )٣(‏ عدو اج ب کیل وگی ء لوالا 

پچ رم م وار سے ایک قول پروی ےک کو ڑی کے دود سے بال موی شراب علا ل س ہے »یوت دود مگوشت 
سے پیا وتا ہے اورکھوڑ بی کاگوشت ترامم ہے لپا ا کا دوو اور دودھ سے بی موی شرا بھی حرام موی ہکان اس ایل می ںبھی 
عام اشا کاقول بر ےک کھوڑی یکا ر ل 0 رم ا ب بھی علا ہے اورامام اشم ویو کا ا سے 
ا نے تیا کر ناورس ت یں ہے یوگ وش تک یکرامہت اک وچ سے ےکر اکر ت مکوش تکومہاح ارد ےو کے 
لیک امیس ز کر ےکی ےکی کے اور اس رح ا نکی تع داداوزٴل یں کی اتکی ی ےا و از ل ا 
اکھوڑی امک وج ےکیوللہ وہ چیا دک زریجہ ےء ا کا کوش کروم ے اور چوک دودے ڈل زوا ان سے بک اطیاءکی 
صراحت کے مطا بی دود ی نڈکالناکھوڑہی کے لے انقصان دہ ہے؛ ای ل ےوش تک یکراہت اس کے ددد ےک طرف تح ری ہیں موی 
اوررورے ومایتخذ من دولوں لال ءطیپ اور پاکٹزوہوں کت 


قال سر و شر نو رت آي عة واي 


ھ70 ان ہے ۔ Oa‏ 


وابي يوسفَ اة ء »> وقال محمد ااي مالك 7 وَالکَافی نان بحل بالِبْقاق, وَعَن 


.ہہ ص ر رو یں سے میم دو کی سے اہ 


محمد د یڈ مدل فَوْلهھمَا ونه اه گرة ذلك وَعَنه اله رقف فِله. 
تر چه: ف مان ہی ںک خر ورلو جب پچاد گیا یبا ںب کا کا دوک تفم ہوگیا او بصرف ایک نت باتی ر گیا تو وہ علال 


تر ستہ 


ےار یز ہوکیا ہواور مھ حرا تین پا کے یہاں اما مد امام ما تک اددامام شای بل فر ہے ہی کرام ہے اور 
ہے اختلاف ا صورت یل ہے جب ہے والا ای سے قوت اک کہ نے کا اراد ہک ےکی اکر اس نے اہو واح بکا اراو کیا تو 


7 ہوا و نت 
الا ظا علا لک ےا مھ وای ے حرا دن ےتا کے تو لکی ط رع معقول ہے دوسری روایت تقول ےک لوان نے . 
اےگرو ھا ہے یس ری بد ےک اکھوں نے اس عل میں نوف کیا لمت 
کے ہوے انور کے شلث (۱/۳) شی ر ےکاعم: 

صاح پ کاب نے بای میل ہے وعد ہکیا تیک ہآ تیرو چ لکر شل ت شی گم یا کر سس کے چنا چ ہا وعدرے کے 
ملاب ھوں نے یہاں ما یی کم بیان فرمایا سے جس کا حصل مہ ےک اکر انور کے بے رکو با کی اور تن ایاگ اکا کا 
رومت ت ہوک رصرف ایک لمت با رگ رات یں تا کے یہاں دوعلا ل اورمباحع ہے ار چراس ٹیل تی اورقازت 
1 می ہی کان امام شحرء امام ما تک اورامام شای یم کے یہاں وہ رام اور ناج ے٠٭“‏ نب اخلاف ال مورت ٹل ے جب 
ا ے ق٥ت‏ ما کر کے ہے پیا ا کے لیے اسے پک تے با لا شات ورام اور ناا ت موی اور 
ات ان جب بی تقو ی اے یا جائے تذ امام تد بل سے می تین روایات اور مروگ ہیں (ا) حراس یرن پت کی 
طرع ان کے بیہا ںی علال ہے(٣‏ )روہ ہے (۳) الشد جا ےکیا ہے۔ 


عوی عے ہے تو ےت اد عو ہد 7ا2 ای راہ وہ رظ ھا PN ESR RPE‏ 
هم في بات الْحْرْمَة فو عليه الام کل مسر خم وقوله ‏ عليه السّلام مااسگر کثیره فقليله 


5 


ر رہ ر سے 5 ہے لے ٤ک‏ دی 7ہ یں ا 2 ا ہرک ىج دود رر وڈ 7ھ سی 
سو ی عليه السلام ماأسكر الجرة منه فَالْجَرَعَة منه خرامء ولان اله لمسكر يفسد ا عقا 
بس دے بر ے دئی سے 99ل ے گے ر O0.‏ ْر 37 7 و سے گڈ دھ ر5 سر و 3 7 
فیکونَ خراما قليله وکثیرۃ کالخمرء وَلھما قوله عليه السلام ((حرمَت الخمر لعينها ويروي بعينها 


ا هواسر ن ل شراب حص المُسکربِالَخریٔم في عَْر الم الف مايره 


.- ٹو دسو عے۔ ووا کے وھ SEPT‏ 


سر و ص رو و e‏ ?ےت ر ر ص پک بر پ3 - 7> ٦‏ 
ولان المفية هو ادح المسكر وهو خرام عندناء وَإِنما يحرم القليل منه لان يدعو لرفته وَلطافته إلى 


ور بوت ویر ر دوعا و ہے روو ورور ۔ث ,چ ر رل ار دو جج 
الكفير قاعطي حكمَهء والمعلث لِعَلظه لایدعو وَھُو في تفه غذاء فقي عَلَی الإبَاحَةء وَالحديث الاول 


چه: رم کب تکرنے کے لیے امام شاق وڈ وغی روکی دی لآ پٹ کا یفرمان ےہ کر راوآ پا کا ہے 
ارشا رکا یکی ےکی ر کر ہوا س کل حرام سے اور پا سے مرو ہے ”نس شرا بک ای گی ڑا کر ہن ا یک 
ایکون بھی رام ے'اوراس لیک سکرعق لکوفا سدکرد ا ےےل رارک ط ررح ام کال وکی رس برام ہوگا۔ 

حا کین ےتا کی دی لآ نف کا ار شاکرا بی ےرام لعیدہ ہے اور ایک روابیت میں اتیتہا روک ہے ان کا 
بل وک رام ہے اور جرشرا ب کاک رترام ےآ پ تاا ےر کے علاوہ میں سک رکوف می کے اتی فا کیا ہے کیو طف 
۱ مغامیت کے لے ہوتا جاورا ل مشروہ پیالہ ج ور ے اوردہجمارے ہاں رام سے اوش اتیل اس وچہےۃ7ام 
ہ ےکیوکم وہ انی رقت اور لطاف تکی وج ےک کی طرف دای ہوا ہے ابا اس ت ےکی م ے لیا اورمشلث اہی کاڈ ہے نکی 


مدع ے ےر س 
غیر ثابټ على ما بیناہ 


3 ہے جلر(م) LLDPE‏ ب دی ایا کے مان یس جا 
وج سے دای یں موت اور روہ بات خود تزا اپا اہاحت پہ بای د ن گا اور کی حد بیث ثابت ت یں ہے جی اکم بیان 
کمچ یں رو خری پیا کول ہے ا لک دی تقیقت مک ہے۔ 

خریج: 


0 تقدمہ تخریجہ تحت حدیث رقم:٦۔‏ 


©0 اخرجہ نسائی فی مکتاب الاشربۃ باب تحریم کل شراب» حدیث رقم: .٦٥٥٥‏ 

© هندہ روایۃ غریبۃ ولکن یرویٰ معناہ فی حدیث عائشۃ الذی اخرجہ ابوداؤد فی کتاب الاشربۃ باب ما 
جاء فی السکر: حدیث رقم: .۳٦۸۷‏ 

0 اخرجہ النسائی فی السنن الکبری؛ حدیث رقم: .١٦١۹۳‏ 

کور و شروب میں اختلاف اورولائل: 

امام شای ایور وشل تی رو شل تت یکوترا مگ ردان ہیں اور تر کم برا ن خر و وہر کیا ے۔ 

(ا جس می کی عد یٹ ہے کل مسکر خم رک کشر چ او انیل وک رسب ترام ے یڑا رتیل رار 
تام ہوگا خواہ وہ شل “ی ہو یا ری _ 

(۴) دوسریی وم لک پاک برفرمان سے ما أسکر کثیرہ فقلیله حرام ن شرا بکی مق را رک سر ہوا ںکی 
مرا رووا ار و ری دای ہوگی اور تچ اسان حرام خوری یس بتلا وچا ےگا اورحعی ٤‏ اورک سر سے اور 
ترام ہے انا کال سک اورترام ہوگا۔ 

(r)‏ تی ری رمل ہے عد یٹ ے ماأسكر الجرة منه فالجرعة منه حرام ن جس راب کا موی کر ہو ا کا ایک 
موت بھی ترام ےا کا ط رز اتلدلا ل حمق ا فی کی طرح سے۔ 

ل دمل بی ےکس راورنشآ ور نف لکوفا س کرو ین سے اپا مس طرح تمر مسقل ہوتی ے اورا اتیل وی رترام 
ہوتا اک ط رح سک رکا کیل وکرم وک کیک ارتل کے جوانے سے ساد ؿھ می لعما کلت اور کے ہے۔ 

ولھما الخ حضرات “ین پوو کی دمل برحدیث ے حرمت الخمر لعینھا قلیھا و کٹیرھاء والسکر من کل 
شراب مجن رراملعییہ ہے اور کال وکی رسب ترام ہے اور ہرش را ب کا کر امم ےہ اس حدبیث سے الع حرا کا امن لال 
ال لور بر ےکآ ملف نے والسکر من کل شرا بکو حرمت الخمر عط فکیا ے اورعطف ما تک تا ضاکرتا سے 
اذامف پا کا مطلب بے ہہ وگ اکٹ رف مرا م ھی سے اور ر کے علادہ دن شراب اس وت حرام ہو ںگی جب و دس ہو اض ءلپزا 
شل کی ج بت سکیس موی ای وقت تک ترام یں مر 

ولأن الخ ان حضرا یک شل وی ی سک جب حدیٹ پاک سے ی بات غیت بی یکف الس انرام ےت 
پر رمت کان اس جام اورپ پیانے سے موک ں س ےکر اورنشہ پیا ہو چنا ار یکو پان پیالوں سے شا ج مونو ایترانی پار 


سابل ER POR‏ ہے الاش ےمان مج 
پالے اس کے لے علال نہوں کے او رآ شر پیالرترام ہوگا ای ےرم تحلق ہوک کوک ننس چ یش سی عل تک یکی یں 
مون یں ا میم مض ان رکی طر ف شوب ہو ہے او رو رت سیل لت مت شرا بک و کر ے اور رآخری پاے ہے 
حائل ہوگاء اہن عھمحرم ت کی ایآ ری پیا نے سے تلق ہوگا اور مار ے کی علی الا طاق شل ت ٹیک ورا مکنا ورس یں 
ہوگا۔ 
ہت وانمایحرم الخ ا ںکا عل بی ےک یگ رکوتا قرا ارد ین خیرفم مل ہے یفخ میں قش لبھی رام ہے الاک وہس 
ٹیس ہوح اورقرشمل کے رام ہو ن کی دہ س کد وہای رقت ادر لطا تکی وج ےکی رک طرف دای اورا یکا کرک موتا ے:لپنرا 
وگ مکش رکا ے وئی ا کا بھی ہوگا اودر کی مقدا رک رترام ہے انس کی مٹرام کی ترام وی اس کے برخلاف شای کا 
ستل ےلو چوک خل ثگاڈی ہہولی سے اورا سکا لم لک ر کی طرف دا یں وج پھر شل درتقیقت فام ے اورنمذراء ٹیل اباحت 
ال ہے اس لے ج بکک ثلث سک رکٹ پیا ہوگا ال وق تک دہ انی اکل سی اباحت پر برقرار ر ےکی ءال سکر کے بعد 
عرام ہو جا ۓےگی ین سر اورت کے لت رق اترام ق ارد ینا برجم ہے۔ 
ام شاق وو کی محل مد یو لک جحاب: 

والحدیث الاول الخ صاحپ برا یدامام شاق ول دغیرہ گی یی لکردہ اماد کا جواب دیے ہے فرماتے ہی ںکہان 
یش سے بی مدب ثآ بے ابت نجس ے؛ چنا خسان نے ای ملع یکرت ہو ے کاک لم اجدہ فی 
شی من کتب الحديت نی بے می کی نکی ںکی. ححفرت ابرائی تی سے مرو سے مايرويه الناس عن البی فال 
کل مسکر حرام خطا ینیل سک رما مکی روات فاط سے او رآ پ فا سے خاب ت یں ے» وکذا مایرویه الناس عنه 
مااسکر کفیرہ فقلیله حرام لم يشت عن البی طا ن ان ترا کی چ کردم دسر رواے کی1 پا ے ابت 
نیس ہےءابذاجب اماد ٹپ کے ایت ای ہیں ت پک یں ےک امت لا لکرنابھی درست اتیل ہے او راگ م ہے 
ل مکی سک آ پا ہے ان اماد ٹکا شوت ےت بھی ان ےکی الاطلاق شا ی وخیرہکی عبت ماب تنس مون ۰ 
ریات یجن غ ری پیا سے پول مو ںگی او رآ غ ری پیا سک ہوتا سےاورصح کی رمت کے بھ بھی اتی ہیں۔ 

صاحب منابہ ن ‏ ےککھا کہ جب آ پا نے می فرمایا کل مسکر حرام تو ع کی گیا یا رسول الله ان هذا 
الشراب اذا أكثر نا منه سكرنا نی اے اللہ کے نی جب تم بی شراب زیادہمقدارمٹش ہے ہی ںبھی نشہآتا سے قال لیس 
كذلك اذا شرب تسعة فلم یسکر فلابأس به وإذا شرب العاشر فسکر فذلك حرام “ نی یکل سک رتا مات ملق 
یس ہے یکاک رکو فو پیا سے پیے اور اسے نشہ ہآ ےکوی حرج یں ہے اور جب دسوال پیالہ ا یکر م موی ہو جا اورنشہ 
آجاے و ترام ہے اس وضاحت سے دو دوچا رکی ط رع ہے بات عیاں مو یکل سک رک ایک مک نیس ہے بل تد اخ راور 
شراب ار کے اق تحلقی ےن نس پیا لے اد شرب سے نش ہآ ےگا ای ےرم تاق ہو (بنا ا /۴۴م) 


دو 


پر 2 ہے ا و و ا و ا 27 E,‏ و 
الذي يصب عليه لاء عد اقب نه باطخ تی يرق َه بع بخ عة حه حم لمَقلثٰء ان 


7 آنٴا ہی لر .2و ھی ےھر سے والی اشیاء کے ان ں ۹ 


ا ۳ رج 74 
صب الْمَاء ريده إل ضعفاء Es‏ غا الكليء لان 
2 و ي 


الما نذا رلا للطافته او ب يذهب منھما قلایہ الذاقت ال فا العب 
ر ن الداهب ء العنب 


زچه: TY yy‏ دہ ی ہوگئی مور 
اسے یدیا چا ےت ا کا م شلث کےع مکی ط ررح ہےاس لی کہ پالی ڈالنااس می خصعف کی یڈ صا ےگاء برغلا ف اس صورت کے 
جب کر پہ ای ڈالاگیاہوادراے انتا گیا ہوک لے شی سے دول وکیا ہوہ اس لیےکمہ پا فی کله انی اطا تک دج سے 
م ہوگا ان دوفنوں میں ےم موگا لپت ہو نے والا اکور ووس ث یں ہوگا_ 
ا شر ےکا 2 

صوررت متلہ ىہ ےک ہاگ ر حعی وکوا ا ای کی کا کا دوت ہوکیا ادرصرف ای ک تلت باق د گیا چھراس ٹل می 
پان لاکراسے پلک یاگیا اور دو ہار ہی گی توا ا کم شاف کے مکی طرح ےن حطر ا تین ےتا کے ییہاں اسے پیا علال 
اور ہا ا ہے کیوگلہ شلت مل ای ملانے سے اس یش زیر رقت اور پچلا بن پرا ہوگا اور جب ال شلث لال چت مرل 
لال ہوئی شات یرت وی طال موی _ 

صاحب بنایہ نےککھا ےک اس طرع کی شرا بکوشراب بو اور شراب مقو کہا چا کوک امام ابو لوست وخی 
برت بی راب استعا لکرتے اور سے سے لوکوں نے اس شرا ب یری ( ید تایآ د یک طر ف مفسو بک ر کے )کہا ے 
اوت دوسروں نے اسے شراب ہو ر کہا ےکا م الا کی طرفو بک کے (بنااا/ -۴) 

اس کے برخلاف ارحص ر۶ اکور میس پان بلاک اسے پیا گیا اورپ راس ٹیس سے دول ج کرت ہوا اور ایی ل بات رپ تو 
وہ شل ثنڑیں ہوگا اورا کا پا کی علا ل یں ہوگا ءکیوکنہ جب حعیر ٤‏ عنب میس ب نی لای گیا و تلا پر س ےک جومقداد جج گی اس یل 
انی بھی بہوگا او رمع رو کنب کا دولل تم ہیں موی راس س ےگ تم ہوگا اور شی مظرارشلث ر ارات 00 
علا لئ ے۔ 


زاڑ می لی گتار بک بای کنو ھی روز ن ی عة ہرعن 
حل مالم يذهب تاه ب م راص لذن العصير قائم فيه من عير غر تر قَصَارَ ما بَعْد الْعَصر . 
تر چه: رار کو روچو ںکانوں پیا گیا چھرا سے پچ وڈ امیا امام ابوعیفہ دای ے مر وک یک رایت کے مطا بن ہکا ہاب کے پے 
اتغا کیا جا ےگ اور امام صاحب سے دوس کی ردایت ہے س کہ جب کک با سے اک دول ضحم تہ ہوجاۓ اس ونت تک وہ 
علا ل کی ہوگااور مکی ا سے × یوت انور عع رآ کے اخ رمو جود ہے جلی اک بوڈ کے کے بعد۔ 
اللغاث: 

يصب 4 انڈیلناء ڈالناء ملانا۔ باطخ 4 پئ کر مکرنا۔ طبخ ایک دف کا پا [المدلت 4 (٣/۱)۔‏ 


01 انال جلرڑما ا بی سو تپ جو ہے دای اشیاء کے یا شش مم 
لإلطافد) بابک یلا چن »رت 
کک مو او دک شراب : اورک شرا اب: 

مورت ستل ہے س ےک ہاگ رشیر ٤ا‏ ر کے با ود اکور یکو 4 ا رب اکر اس وڈ گی تو اس کے استتم ا ل کاک م 
ہے؟ اس سال میس ا مام وش سے ددردات یں مرو ہیں۔ 

(1) کی رایت ون :کیاکی ہے بی سپ ہکا لک علت کے یرف پک سای کال چ اور یاد میگ پچان ےکی ۱ 
ضرورت نیل ے۔ ۱ 

(۲ دو ری رایت کہ کان کے بعد ج تک ا کاو یس ہیاس دات کک دو لی با ,2 ۱ 
تر کے بفی بھی اس میں عصیرموجود سے پا نچوڑنے کے بح رک طرع ہوگیا ن جس ط رع ععیر وت 
اتا ا و ےر اغ کرے۔ 


>5 9 7 دو اد ردے 1 3 : َ‫ ر او 3 کادے 2 س۔ 
ولو جيع في الیٔخ التب وَالمْر أو بين الم والزبیب پیل تی يذهب ا لن المْرَإِنْ گان 
ق 


یکتفی فيه بأذئی َة فَعَصِیْر التب لبد ا کک یب نې خی رق ی 


رجه یدڈوڈسا سی سر میں مع کیا گیا تو ج بتک ا کا دوش نہیں موک eT‏ 
یں ہوگا :اس لیک امہ چت رس پلکا سا ہیا نے بے اکتا ءکرلیا جانا ےکن جب صحفب کے دولل کاضم ہونا ضرو ری ےا اطا 
اس می بھی او ری جان بک اتپا رکیا گیا سے اور ا ہے بی جب ععیر ٤‏ اکور او رش تم کو کیا جائۓے ال کلک وجیسے ج ہم مان 
کے ہیں۔ 
اللات: ۱ 
طبخ 4 پان۔ لب پ ور الزبیب شر _ 
اکور کے اتکور وغیر ولاک ہا ے: 

وریت ستل یہ ےک اگ راو اورت رکوہ لاک یا عدب او رکش کا لاک بی گیا تق ج بتک ا ںکا دن ٹن نیس مو ال دثت 
تک اس میں عل تنج ںآ ت ۓےگیءاس ل ےک گر چت یٹس پا سا پچانے پر اکنذاءک لیا جاتا سے او رس ولی پیا نے سے اس میں عات 
ہا ےکن چوککہ یہاں اے اگور کے اتیک کی کی چا لیے اعقیاطا ہا پ حن باو یچ موی اور چون عع عب ار دو 
لث سے ہو علا ل یں ہوتء اہراج بتک عنب اورت ر کے مو ےکا دولل م شس ہگ اس وق کک اس می ںبھی حلت 
ںآ گی۔ 

عم ر عب او ریت رکابھی ےن اس خلیط بھی جب کک دون ہیں ہوگا اس وف ت تک علت یس پا موک _ 


ٰ0 ہے جلرنما۔ FIER‏ تھی یب سے وای اشیا نک بیان یش ۲ 


ےو ل و 


لو طب َع الم وَالرَیْبِ ای طحو م اع فی تمر و رب رن گان مَاالكَع فيه َا يرا نت 


SG EE 


سے۲ 


و ہے ےو 22 وو 


ء والمعنى تغلیب ج جهة الحرمَة. 
تڑچه: اور ارت تمر اور زی بک باع ایا گیا راس مل تم اش ڈالد گت ارا یس ڈاٹی جانے وا ی مق رارک مول 
ےس ری ھی سس 4 
مہو میس تق کا ایک پیالہڈالد گیا ہواورسبب جہت 7م وغل د ینا ے۔ 


تنحخ: 


ریت و رق دی کے ل ی ات ن ر ات 
ڈالد ایت ید میکھا جات گا کہ ڈالی جانے وا لتر از ریبک س مقدارش سے اگر وہ اتی قدا رس م وکر ای سے نیہ نہ ا جال ہو 
یی مول ہو کو تر ٹنیس ےپ سا علال رسکی اور اکر یاد مقار میس ڈا یکی ہواورا نشی مقار ے نمی نا 
انی ہو رتچ مطبو خغ کی جوحلم تھی و ہمت میں تبد ہل ہو جا ۓگی اورج سط عویزمطبوغ مس ایک پیانشی تمر ڈالدک جائے نر 
ا کی عل ت قرمت سے بدل چان ہے اک ط رح صورت تلہم بھی کور ہف رام مو چا سے کی »یوگ ضا یہ س ےک جب مال 
وتا مک اجا ہوتا ےلو جااب حم تک بی دی جال ے۔ 


ولح في شربه ل لان الحرم لو حياط وهر في ال یی زه زرل خوت عن 


يذهب ناه لم يَحلّء لان الْحَرْمَة قد تَقَرّرّتُ فل ترتع با چ 
ترچ : اوراسے زین یں مک ہے ؛کیک تم اتید ےک ترچ ادر مدش ات (حدکو)ش مکرنے می بی اعقیاط ہے 
او راگ اشمید او کے بعدٹمر ور ہکو ایا گیا ہا لج کک اس کے دو ٹنم ہو کے تو بھی دو علا نیش موی ءاش لی ےک حرفت ابت 


ات 


ہیی لہا پچانے سے و یں گی ۔ 
و 

ا ے می کہ بے کے بورح رت ر می ل تم گظرو eS O‏ اول 
تس اس لی لا ےنس برع جار مرل کیو کیا عداو ای کے وجوب کے لیے دودو چا رک ط رع ج مکا ۶ ہونا 
ضرورکی ہے اوراحقیاط وا لے کک ٹس احیاط کی ےکہعدکوساق کرد یا جا ال لے اس صورت میں مد پار ی یں موی ۔ 

ولو طبخ الخ فا چ اھر ق رہ ا سے لے غاب ہوں سن جو زک اد راگ ویر سے پچ ہوں 
اور یں پکادیا جا ذ ای کیل سومرہ بے سے ان یش صلی ںآ ےکی اور پھر جب ان رمت ثابت اور راع o‏ 


7 ہے بجرم) - EOE OF‏ ئے وای اشیاء کے بیان میس 4 
یا چا سے سے دمت اور زا یس موی وی سے 
قال وَلااسَ ااذ في الاو وَالْحَشم لْمرلبٍ رن لہ عليه الام في حي فيه طول بع کر هذه 
الأرعية قَاشْریوا في كل كرفي قان ارق لديل شيا ولحرم ولاتشربوا لكر رک ذلك بَعْدَ 
ماخر عَن النهّي عَنه فَگانَ تاعا له. 

ر چه: مات ہی ں “کرو کے مرتی میس ہر ری کی ھل یں اورہارکول کے ریک سے کے ہوہے ٹن یی خی بناے می او 
رن نیس ہہ اس ےکآ پ ہے ایک طول حد یت مم ان تو کو بیا نک نے کے بحدفرمایالکہ ہشن یش ہی کک تن 
دک چ رعا ل رتا ہے اود در یی ہچ کوترا مکرتا ے اور کر نہ ہآ پ کے ہے جملرالن بتقول ےش کر نے کے احفر ای تی 
BA‏ یا ۱ 


لیر 
س 


9 اخرجہ مسلم فی كتاب الأشربۃ باب الٹھی عن الانتباذ فی ق :£ 

پچ یی برتوں میں نیز مھا ےک 

کے ہیں اور تا کول ی ای شی ایک پا کا م زفت ہے :شس رشن پر دہ اٹ لگادی چان ہے اسے مز ت کیچ ہیں عبار میں 
یا ن کرد سک اکل ےس کڈ مان ایت ٹ دراء ویر نائی بتوں ش شر ب بای باک کین جب شرا بک مت ازل 
و 5 آ پ ہک کن کے مہات لوگو ںکو ای سے فر ایا یہاں ک ےک رن برتتوں میں شراب بای ہا تھی یں کی مو 
ااستعال تر اردیاء اور جب دترے در ےلوگ شرا بکواورش را اپ کے تتو ںک ومول کے نو ٣‏ رتو تما لے o!‏ 
اوراپا دتگودکرآکی ءال عبارت میس بی وضاحت سک دبا ہعتم اور رت وغیرہ نا می ہتتوں میس خی بنانے سکول حرج نہیں 
ہے کیو ارشاو وی سے فاشر ہوا في کل ظرف ین رط رح کے تن می سکھاڈء چیہ ای سل کہ می دا سی چ لوطا لک ے ۱ 
اورت تی ترام ادرا پ ہے فاشرہوا فی کل ظرف کا بجملہ چوتک دباء وغیرہ کے استتعال سے کرنے کے بحدفر مایا سے ای 
لیے رف ما ای ابم کے لیے نا وک ادردباء ہعتم یرہ می سکھانے ؛ پٹ کی عل ت ہو دک رآ ےکی _ 


اکسا شس 9 ر _ھ۔ جھ ود_ کر 7ے دو روو ےت 


انما يد لہ بعد تطْهيره قان گان الوعاء ييا عْسَل ف قیطھر وان گان جَدِیدا طهر عند محمد 


ايه عرب الْکمر فيه بعلافِ ال تی بي وعنڌ ابي يومف ايه يفف في کل مرق رهي مسئلة 


4 


يدر بالعَصرء لٹ عن ایی عیلقة لی مھا ما ةبه ای ی رکا خر ج اما ضا کل 


و ووو ا 
سیر بحگم بهار 


7 اکا جلرزڑم) مد ہر OER‏ نے دای اشیاء کے بیان یں ۹ 
تنجچهہ : اوران رتو کو پا کر نے کے بععدان میس نیز ہنائی جات ےگا راہ بین برانا ہو تحان مرح دھویا ہا سے تر یک 
بوا ےگ اور اکر نیا ہو اما مم ہا کے lb‏ کے یہاں پا کی ہوک وکا لن جب ہویچگی ہے٤‏ برخحلاف پرانے بین کے اور امام 
ال ولوف وٹین کے رت نت ون رت ات 

۱ قول یر ےکہامام ابو لوست وی کے یہاں کے بعد وکر ے پا ی مرا جائۓے جیوٹ جو 
ق بر نکی طہار تک نیمک دیا جا ۓےگا۔ 
اللاث: ۱ 
ل الانتباذ نیڈ بنانا۔ الدبآء کد وکا مرن طحندم غا ہم یکا تی۔ امز قت ی بن پتارکول ور سے 
پش کرو ای ہو۔ إععیقًا ) اء بوسیدہ اتجفیف پچ تن گکرنا۔ انعصار 4 گڑنا۔ 
مور ہپالا بر وں کی مار تکا طر 2 

صو رر متلہ ہے س ےک دبا اورم وغیرہ نا می جو بر چیہ سے نا پاک تے اب اگ یں استعا لکیا ہا سے اوران یش نیز 
وقیر: رنائی جا تو لی تن مرتبہ دعویا جا اور یجان مرجب وتوا ان کے لیے طہارت اود ایی سے“ یئ 
بین اک ہو چا تن از اکر یی نیا ہو اما مرحم ول پچ کے یہاں ای کک اکر طر بیقہ ی ہیں ےکرک اس می شراب او 
ا ہیں پرا ا بت کو ککرن ےک یکوی داوگیں ہے امام ابو یسف وای فرماتے ہی ںکہ سے 7 


پا کک نے کے دوطر لے ہیں ۔ 
(۱)ا سے تن مرتبہ دجو یا جاۓ ادد ہر پم رجہ اسای جاتۓ جیسے نہ وڈ ی جانے والی کا ب یم س کراس ےکک مہ 
مکھایاجااے۔ 


(۴) دوسراعلرییقہ یہ ست ہک ای بیشن می بای تل رگ ر کےگرایا جاۓے اوران دف گر ایا جا ےکہ ہشن ہوجات ےکہاب ال 
ا ی چ کا یں سے تب دو یا اک بدجائےگااوراس کے استعا لکی اچازت ہوگی- 
ا او یشيۂ و برح فِبهَاء وَلَايكرَهُ تَخِْیْلفَاء وَقَال 
الافيي تايه يكره التخليل ولايجل العَلٌ الْعَاصٍل به ان گان التخليل يالقاءِ شَىو فيه قول وَاجذاء 
رين گان بير اء قي ءي تل فی ال لايل ۾ کر أن يي اشغ یراون ار على وج 
التمَولء رالامر بالا تاب اف رت ل9 عليه السلام نعم الام لعل رن بالتَحِلیْلٍ رول 
الف المَفید وب صِفة سی حي سكين الضَفٰرَآء وسر الحْهٰوَ الذي بہ وَالإصلاح 


لہ ئخ رےھ 


مباح» وکذا الالح ِلمعَالح اعارا باشل ؛ بنفسه ۾ وَالباغء وَالاقْترَاب لاعدام اقساد فَاشْبة الإراقة 


ہے دالی اشیاء کے میا میں ٠‏ 


ج آفادء YEO‏ سن 
َلخلیْلاوْلي لما يہ مِنْإِحْرَاز مال ِي حل في الثاني تاره من ابل به. 
کچھ : کے می ںک نرحب مرک م کی ت علال موی خواہ بات ودود رکب کی مو یا اس می سی نز کے ڈاے سے بی ہو 
اور اسے سرک بنا کرو و یں ہےء امام شاف وا رما تے ہی سکس کہ نا اکر دہ ہے اور سے بنا ہوا مرک صلا نہیں ہے اگ اس میں 
کوئی نز ڈا لک سرک بنا گیا ہو اود ایک بی قول ہے او راگ راس می لکوئی چ ڈانے ایر کہ بنا ہو اس سرک ے تحلق امام شاپ 
لپ کے دوقول ہیں ءا نکی دمک یے س کہ کہ بنا کے مم نر سے بطر ول خزد کی اختیا کر نا ہے حالانک شراب سے بک گم 
اقتراب ےمان ے۔ ۱ ٠‏ ) 
مارک دی لآ پ نف کا یہ ارشا کرای س کہ سرک “اق رہن سان سے اوراس کک کرک ونانے سے وصبِ فر زال 
جا تا ہے اوور کا وف ثابت ہو چا تا ہسے یی صفرا او کن د ینا ہو کوت ٹا اس کے ذ ر پیا کر اورعضہ کی اصلان ' 
کنا مباح ے یز انس ری اصلا کی مہا ہے ج کو ں ٹک مآ کے اوراے پات خو رک نے اورد باغشت د ے رال 
کیا گیا اور ای سے قر مت فادکو زا لک نے کے لیے سلپ ایا کد بہانے کے مشاہ ہو اورشرا بکا کہ اتا اوی سے اس 
لی کرای میس ایی ما کا ا از ے جآ یرہ ز مانے یس علال ہو جات ۓےگاء لپا سرک بنا ےو و وش اتتا رک ے جواس می بتلا ہوا 
بت 
اللغاث: 
تخل ) رہن ہاا۔ ہلل مرک والح :ان ب حول پہ مال نان ال قراردیا۔ لادا 
ا ہرد 2 او ا جاے۔ افر آء انان تم یس اخلاط ارہ ٹیل سے ایک ظط پت ز ہر پلا مادہ- 
التق ڈیٰ )نزام لکرنا۔ الا راق بباد ینا ضا عکردہنا۔ الا خر از سیڈناء اکٹھاکرنا۔ 
9 اخرجہ مسلم فی کتاب الاشربۃ باب فضیلہ الخلء حدیث رقم: .۱٦۷‏ 
شرا بک کے میں تپ کر ےکا عم اور اخاف: : 
مورت متلہ ے ےک جار ے ہا ل رکا رک با کی ال ے اور ازو رک سرک بن بھی علال ے اوران سلوی 
قاصت او کہا ہت کل ےا کے برخلاف امام شای وی کا ملک کر ری مطا کروم ےب رارت رلو چ 
ڈا لکرسرکہ ہنا یا گیا تہ وہ علا ل کی ہے اور اگ کو نز ڈانے !خر رکا مرک بنااگیا ہو اس می امام شاق وھ کے دوقول ہیں: ٠‏ 
( علال ہے (۴) علا لی ےء ا نکی دی ہہ کر رآ کرم نے خر سے تی اوراس سے ایا بکر نے کاعکم دیا ہے اور ٠‏ 
اہر ےک رکا مرک منانے می اس سے قریت بڑھانا ہے اورا کا کک نا سے اور اباب اور ار اب مع کھطا ناد سے اس 
لی رکا مرک انا علا لاک ہے۔ ۱ 


3 ہے بلر) LE POR‏ ہے دا اء کے ان می جا 

ولناالخ مارک دک ل ہے ےکآ پ ہے نعم الادام الح ر اک ر کک کیت رین سا ن قر ار دیا ے اور چوک شل تاور 
تل ف رکو فی لیس بیا نکی ہے اس لے ررر کا سرک عطال ارما ہوگاءاو رض ت رکے ما ہو ےکی تی وکل یہ سے 
کہ کرک بنا نے سے ترش جو فاسد مادے ہو سے ہیں وہ ال موچ کے ہیں اور ای سرکہ سے اناف اعضا رعش صفرا کسی ن تی ے۔ 
شہو نتم ہوئی ہے اور انا کوخڈاء ۲ ہے اوتام ر ےک شد چک اصلاں مہا ہے اس لے ای توا سے سے غر ی لیل بین 
اسے سسرکہ ہنا کک مہاں سب یوک سرک کے بنانے سے دہ دی رمصماغ کے لی ےبھی کا م1 کنا سے لپا جس ط رح بذ ات تو دخ رکا 
سرک بن جانا علا ہے اورمردار کے پچھڈز ےکود پا غت د ےک رکا رآ مہ بنا نا علالیٰ ے اک ط رع ش رکوس کہ بن اک کار مہ بنا نا کی لال 
اور چا ے۔ 

والافتراب الخ یہاں سے امام شاق وی کی دی ل کا جواب دیامگیا ےج کا ل بی کہ ا با لیر ے 
ی ںکیش رکوس کہ منانے ای سے تر ہت بھی ےمان بیترت ای کے فسا وو مر نے کے ییے ہے اورق رآ نکر کم نے اس طرحع 
کیاقریتہ سے تی لکیاہے تی گیگ اور برانے کے لیکو ٹس اس سےقرہت افقیارکرےفے اہر ےک بیقرب تچ 
ہوگی اہی ط رح صورت لہس اسے سرک بنانے کے لی بھی اقاب ی موک اور رآ کرم نے جس اقتراب سے کیا ے وہ 
وی اورپ دالا اقتراب ہے اور کی ما نت کےل ‏ بھی قال ہیں ۔ 

والتخلیل الخ ا یکا ماگل ےک یتکور اث یا ہبہ ویره یں شرا ب گی ای کے لیے ای شرا بکوسسرکہ بنانا 
ایے بہانے اور ضا کر ہے سے اولی ادرال ہے کو اکر چ بیشراب ہے اور ام ےکن جب وہ ا سے کے و 7 اترم 
چ لک را یکا سرک نا لگا تو پرا یکی حرمت ملت میں تب ربل جہوجائۓے ےکی ؛ اود ال کا بنا ہوا سرک علال ہوگا ننس سے ا کا ال بھی 


جا گا اورکا مکی یل جات ےگا- ٣‏ 

7 00 ا 
وَقبل ايهر سے SS‏ 
یج دی الال على کا قلا۔ 


جه : اور ج بق رس رک ب کی نو جو بیشن اس کے متنا تھا وو ا ک ہو جات ےگاء د پا بتک بالا حصن : ر 
گئی ہو ایک تول ہے سک ووی جع پاک ٢وا‏ ےگ 0 یں و کک قر ان جب پل 
لہ سے دوو گیا اور وٹ را 011/7 7 مک ےر با الیگ بچھ راس میس رک کر کیا تو میتی 
ن الال اک ہو جا ۓگا لی ناک فقہاء نے فرمایاے۔ 
اللََات: 
طیوَازِیٰ پ14 سے سا ےہ تتقائل متوازکیہ برا بر سرام الاناء) مرن اسب نک ومن ساعة چ اورہء 
ٹور کے تو رأء ای وقت_ صب پچ انڈریلناء خا یکرناء بہاد ینا ۔ 


7 اټ ایا جلر(م) SATO DOO‏ ہے دای اشماج کے بیان نل 1 
سرک بنا جانے کے بعد برو ںکی طہار تک مل : 

مورت ستل ہے س ےک ایک بر ں ش را ابرم SBE‏ چیا حصا کی س کہ کے سا تی تل اور بلا 

ہوا وہ سب پاک ہو جا ےگا کن رت کا اد ری حص جوش راب اورس کہ سے الگ ہوگا دہ پاک ہوگا اک ؟ فر کے ہی سک اس سل 
ایس دوٹول ہیں۔ 

(۱) علا صدراشمید ویر کا قول ےس کہ یئ دانے پاک کے کے تاب موک بی کا دہ حص بھی پاک ہو جات ےگا۔ 

(۴) لیکن دوس راقول ہے س کہ وہ حص پا کک ہوگا ۔کیوتک اس ٹیل پیل شراب ڈا یکی ی اور شراب کے خت اج اء اس 
یش پیست ہو سے ہیں ای لیے لے فادہا ںکک مرک یچ !غیرد« حص با کیل ہوگاء ہاں گر بت کوس کہ سے دو یا گیا اور یمر 
اس میس ڈور نف رآ مرک بی و اب پودا بن پاک ہوجا ےگا کیرک اس کے بالا کے کی مرکم کا سے ایی ہی اگ سی 
ہرک سے شراب أظ بی اور با یگ راس میں رک کر کی تو بھی دہ تی ف الال اورفورأ اک ہو جات ےگا گیگ جب شراب کے 
بح دای بین یل سرک ڈالاگیا فو اب سرکے کے از اء ی اس یس پوو ست ہو کے اور سرک صلل ہے ات “ی پک ہوگا۔ 
ال ويره شرب دروي الکمْرٍ ساط به یہ رن فيه اَجْزَاءٗ الْحمْرء وَالإنيقاع بالْمُحَرّم حرام لھا 


SII‏ 91 کے سیا رص گ5 کے تی 2 Sr‏ و سے 


اجوز ان يداو به جرا ٦‏ ھ9 َلأَن يَسْقَيّ يلاوي ولال على مَنْ 


رر مس ا ب ۔ وصے لور ظ2 دہ وو و 


سَقَاه» وكذّا لايَسّْقيْهَا الذَرَاب» وقيل لا تحمل الخمر ال َا دا قدت إلى لمر لاس به كما في الب 
رالميتةء لاقي الذُردِی فی الل لاپاس به دنه صي حا لیکن اځ حمل الل اله لَاعَكمُة لما فنا . 
تز چه: رام ہے اع سرس رای اک شرا بکی اٹ پیا اورا مر اکرو ہے کیو پٹ میں قر کے 
اقزاء سے ہیں اورترام چ سے اٹھانا رام ہے اسی ےب جائنئیں سے خر ےکی نما عاب ےکر باجائوری پیش کے 
ہو نز کا علا کر ےد یی زگ یکو پلائے اود ضہجی دوا کے یکی ےکو لا اور (اگر لادی )پال اقش پر ہوگا جو 
پلا کے اء اورا کی رح چاو رک وی شراب نہ پلا کے او دگاگیا اک ہائوروں ےی شر ب اٹ یکر نہ نے چا ےکن اکر انوروں 
کو ی ککرشراب کے پا لای ا گیا وکو ی کد ہے جیسے کے ادر مروار یس ادال مرک می شرا بکی ہمت ڈال یکین کوئی مرج 
کل ہے ال لے ےک ہلص کی مرک ہکن چا ےکی اور سرک کو اع فک طرف نے جانا تو باج ہلان اک بک مہا یں ہے۔ 
اللغاث: 


ری الحمر )شراب ل مث ِ7220 ۔ لاتتقا ع فدہ اٹھانا۔ اید اوی علا 
کرن۔ الل سر 


تر رابک درداو ر چٹ کا عم : ۱ 


مورت ستل ہے ےک شرا بک سے تح کیو یھر 


رر نام (Lr ORIN SPIE Se‏ 
کی یٹ می نم رکے ابت اء ہو سے ہیں اورخمرترام ہےءلہنر اس کےکس بھی ج سے اٹھان علا لکد ہوکاء ای لے فتہاء ےکی 
ہ ےکہ نت خر سے انان کے مکا علا کنا درست ہے اور تہ تی جا نو روغ رہ کے ای طرح نہ کی ز کت پاتا رست سے اورنہدی 
تی کو بربناے دواوعلارج خر پل ا درست سے یوگ ا می تم رکے نات اقتراب لاز مآ ہے عا لامک شرت نے سیل ال سے 
امتا بک اعم دیا سے ای اروش چیا جاور کی اورکؤر پاتا ےا ا لکابجرم پلانے دالا وگ اورا کا وبال اک پرھائدہوگا۔ 
وقیل لاتحمل الخ اک عاصل یہ ےکہجانورو ں کور یلا ایا ر ے ا کا علا خکر نان دو رک بات ےھر سے ش لع تکو 

ات فرت س کہ جانوروں کے پا تم راٹھہ نے جانا بھی درست یں سے ہا اکر انورو کو پا ککرتھر کے پا نے جا گی تو 
چ رکون ضر نج ٹنیس ہے کے مردار اور کے کا معاملہ سی ک مروا رکو ای اکر کے کے پا نے انا یں سے پال کک ےکوھردارکی طرف 
کنا اور نات ہے ای رع یبا گی ہے۔ 

بہ ولو القی الخ فرماتے ہی ںک ہاگ ری ن ےکی پم ٹک ورک شی ڈالد یا کوئی فی ہے ای لی ےک جمٹ جب مرک 
نج پڑ ےکی توو وی سرک بن جات ےک لت یر دیان دہ کسر ہکواٹھ ام ھمٹ کے پا کی نے جایا چاتے ت ہک نٹ اٹ کر کہ 
یش ڈالی جا تککہاجقتابگن اھر با ر ے ادراق اب تہ ہونے پائے۔ 
ي ارب الي ن کم گر وکال الشافمي الاب داه شرب جرا ِن 
حمر رلاد ليله يدعو إلى يرم ما في الا بن الوه نة قان اقصًا فَأَشَْة َير لمر ِن 
الأشربةء لحد فا ا۱5 بالشکرء وَل الْعَالبَ عليه لفل قَصَارَ كما اذا عَلَبَ عَليه الَمَاء بالامیرا ج. 
رچه: فرراتے ہی ںکہ مث ہے وا کو عدننی ای جا ۓےگیا گر نش آور نہ ہو امام شای وای فرماتے ا سک پٹ ہے 
وا لے عدا جا ےگیءاس ل ےکا نے شرا بک ج پیا ہہ ھار ی ول ہے ےک چٹ کل اس ےکی رک طرف دا یں 
ہوتا > کوک میت ں میں اس ےنفرت ہے ارامہ ان ق رمو اوشر کے علادہ ارہ کے مشا موی اود ویر اش ر 
ٹیس جاورا ل ےک مت مل نالب ہو چا ایا مکی ت ےک لی ےکی دج تنب پان فا بآ گی ہو_ 
اللات ٠‏ 
الا ع یں فرش ۔ وار ددر ہنا شف پچ پھر جن۔ 

شرا بک پٹ پینے اعدو غ رہ : 

صو ریت سل ہے ےک ہاگ رکون ری پٹ 1 نے مار ے بہاں جب کک ا ےنآ ۓ اس وف ت تک ای صر 

یں مگ ےکی دنین امش فق ہی کے یہاں اس پرحد کے کی خا دنآ سے یآ سے ٢١م‏ مشا وط کی وکل ہے کا ی نے 
ہر کےا اء یش سے ایک جز کو پیا سے اورا سے قھام ۱۱ء کے سات رام ہے اذا یٹ ہے وا لے بھی حد ار ی کی ہا سے 
کی مار ی پیل ی سک پھمٹ اکر چ رکے اب اء یل سے ےکن اس ل قرت ب ہوتی ے اورا ک تمل اس کےکش رک وای 


9 نا بل PFO‏ ےی کر ےد عتشرظہ 
نیس ہوتاکیونک بیو ںکواس ےرت ہے لذا تچ ٹنم ر کے علاد و دیاش بکی رح ے ادر دک اشر ہکا ہے ےکم اکان کے کے 
سے انشآ ہا ےا عد ار ہوگی ورنننیس لپا چام ٹکابھی میں تم موک اک ای کے ہے ےنآ ہا ےو عدواجب موی ور نہ ت 

ولان الغالب الخ جار یکی ول ہے ےک تید ٹن رکی تبہ می ںٹٹھی ہوئی موی سے اور ہک خراب او رئ ریش رای پہ 
الب رک ے لیا رف ل د ی ہے ناب ات پ ےن رین 
نکی ہا چٹ ہے وانے بھی مک کے بفیر میں گےگی۔ 


ويره الإحیقانُ بالْمْر وإفطارها في الإحْلیْلِلَنَه اوناع بالْمُحرّم وجب لحد لدم الشرب وهو 
السَبَبّ» وَلوْجُعل الْحَمْر في مرو لا توگل لها بھاء > ولاح مَالَم گر من نه أصَابة الطبخء 
پ2 رہ اکل خی عجن تا جين برقيام أَجْرَاء امرف 
تزچه: رز ےرت .۔ ناکھردہ ےکک ےترام چڑ سے اقا ہے؛اورحد واج ب یل موی 
ال لی ےک شرب معروم سے چیہ وی وجوپ عدکا سیپ ےء اور اکر شور می تماد یکی تو شود ینوی کھاا جا ےگا کین تھی وج 
سے شور ب تا اک موی اور ج تک ال ن واجب کی انان ب گی سے اورائیی روٹ یکی پاھروم ے 
جن س کا آ ٹاش رےگوندھ امیا ہوء اس ل ےک اس می تم ر کے اجنز ا وموجود ہیں۔ 
اللغاث: ۱ 
ان4 الإقطار چ قطرے بکانا۔ مرق شر إعجین ٦4‏ ا۔ 

شرا بکولطور ملا رج استعا لکرم : 

مورت ہی را سے اڑا سی تکام ے او رورغ الاک والاستعال ےلپ زا تو رک باعلال سے اور تی ال 
سے مق لیا اع سے اور ہنی اسے کر کےسوراغ میں شتا اور ڈالنا درست +0 گے سے ام چچ کے سات نع اٹھانا 
ازم آ تا ہے مالک ام سے اشا ۶ا ادر ئا ےت *م اگ رسی ےر سے صق للا اس اپ ذکہ کے وران 
ڈال لیا تو اس پر انیس جارئی موی کوک و جوب مرکا سب پت ہے اور یہاں پیا معد دم ے_ 

لوجعل الخ ا نے شور می ںتھمرملا لیا تو اب اس کے لیے ای شور کوکھانا جائ یں ع ہے الب اشور ے 
ا ن اد سے شر ےو ر مانا ام سےاوداگ کی ن ےکھا بھی لا و جب تک اسے نشہ دآ ےکی 
اس وف کک اس پرح دیس سک کی یرتک مھا تم رشور ہہ کے ساتھ کی سے اور ول شراب شل دوب مد ےیک شرا 
ہے اس لیے بدو ر ہیں واجب مول _ ۱ 

ویکرہ الخ ات جن 0ھ وک 1 آ ڑا تر کون امیا ہو دا ےکھان کک یردد ے کو روٹی مت کے اجزاء 
بل کے ہیں اور رر چ ہا ں موب ےگ پچ بھی ا کا اسقعال رام نو ہیں کا نکر ورور ہوگا۔ 


AE tt AFL SEO sig 


IT‏ ا 


اس سے پیل یہ با تآ یکی ےک ہاگ رععی رحن بکو پک گیا تو جب ت ا کا دول نیس ہوگا اس وق تکک دو علا ل نیش 


جے جب جھ 


ہوا سس و ناش لے سنا 


ہپ اھ ا 3 سے6 7 وا تر r‏ ہی رو رر رق 0 اة لس 

صل أن مَا ذَهَبَ بغليانہ ب بالنا ر وقذفه بالزبد یحعل کان لم یکن ویعتبر ذِهَاب جک ئن 
میں 7 3 ا رت اا ہے ا ت ١‏ ا عف یس رج 7 e‏ کیا ود2 اش 2 ت 7 سو میں چ 
الباقي» بيانه عشرة دوارق من طبخ فذهب دور بالزبد ي ۳۳ ا ا 
مر 7272 یھ ت کت ۲ و و ہے مر و یی بے و کدے ھے و ا ر و ان کی ص 7 
وقي الغلاث قيحلء لان الذي يذهب رَبَدا الْعَصي او ما يمازجه وایا ماکان جعل كان الفصیر تسعَة 


سے سر ےک 


دورق فیکونَ لها اه 
تنجد: ال ہے س ہک جو مقدا رآ فک وجرسے جو مارنے او رچھاگ مار نے سے ہوجاۓ اسے معدو م شا کیا جا ۓگ اور 
بی کے دول تکام ہون مت رہوگ کلت باقی علال ہو ہا ےا کیل بی کد پیانشیرہ ایا گیا او تاگ مار نے سے 
ایک پام موی بای شی رہکو اتا ایا جات کہ ے پان تم ہو جا یں اورین پیا نے باق رہیں ء لپا وی تین علال موک کیرک جو 
جھاگ ب کم ہوگیادوشیرہ ہے ب ای ےکی ہوگی چ ہے اور وہ جوجھی ہو ہو ں قر ار دیا جات ےک کشر ولو پان تھا اپا ا کا لت 
ین پیا ہوگا۔ 
اللَات: 
لقن یچ جو ما رن أبا لکھانا۔ ال رہد 4 جاک دورق شرا بک ایی پاد 

موس قدا ریک مک جانے کے بعدشیر ہکا علال ہوتا: 

کل عبارت نے جک ہہ بات اد رک کہ دوَارق دور یل ے اور دور شراب کے ان کنا نام ہے عیارت میں 
یا کرو س کا عاصل یہ ہ ےک ہشیر عن بکد پیا ےکی صورت مم لگ سے جو ماد نے او رجاگ کے سے خر کی جومقد اش 
ہوجاۓ اسے اص او رجموگی متت ار ےکم اورمحدروم شا رکیا جات ہے چنا ناک ری آ ری نے یں وار ق شی پھکونے بیس رھک ا 


7 لے بلر) SELLA IER‏ ہے دای اشیاء کے مان مسج 
ار جو مارنے نی زچھاک کے سے اس میس سے ایک دوار یت وکیا تڑاے لو ں کہا جا ےک کہ وہ ایک دورق شر تھا ی یں ا 
اب اق نو دورتی میں سے جب دوق تق دورق رخ سے وا سے اون ددرت ھی کیا ر اد تن رورت مال ہوک 
اورا کا اتال ما ہوگا- 


ات ک9 را ا ا 7 f‏ 

رصل حر أن الْعَصِيْرَ إا صب عليه تا قبل البح د م یع بمائه ِن گان ا ء سرع ذ با لرقته ولطافته 
1 قعم و ب 

بُح الي عد ما َب دار ما صب في ِن امَاءِ حتى يهب اف لان الذاهب 


ہر 


الثاني العصير فلاب من ذقاب لكي العصير . 
ترچه: : اوردوسرکی اگل ہے سب ہک جب شی رہ عد بکو پیا نے سے لے انس میس پان ڈا کیا بم پان کے ساتھ اسے بای کیا تو 
ای انی رتت اور اطاف تکی وج رے پش ہوجائے و اق یکوشیرہوی ڈالے کے پان کی مقدارشم ہونے کے بعد ایا ا جائے یہاں 
9 کے دولل تم موا ںای ل کج بینم موا ےد ہیی ہے اور جو دوکر ےنہر ر ہوا سے دو شیرہ ہے زا ره 
وا عم مون ضروری ے۔ 
شیر سے یس پان ملانے کے بعد پیا کم : 

ہے ہیں شیر نب کے پیا ےکا دوسراعلر یقہ یہ ےک راہ بے سے عله ای مس پان ڈالد یل گیا اور ھر پالی کے شیرہ 
کو پیا گیا اگ بای ایی رتت اود اطاف تکی وج ے جل ری تم ہوگیا تو ھی شر ےلو پھر بکایا جاے بیہا لک کاک ھجب شی ہکا دو 
مث نتم ہوجاے وتک ج چ کی دفعہ بے سے ہہوکی ج دہ پا لپا اس کے ہون ےاکوئی اتپا رننیس ہوگا اس لی 
شیر کی علت کے لے ای کے دول کا بل او رپ یکتم ہونا ضروریی ے۔ 
ران گن دهان ما تغل الْجُمْلَة تى يَذْهَبَ اا بی ها جل ن ذهب النْلَان مَا٤ٗوَعَصِيْراء‏ 


E‏ کے5 وو 


والللت لاقي اء وض لاڈ كما اد صب الْمَاء فيه بعد مَا ذَهَّبَ من العصير بالعلي لَه . 
رچه: اور اکر شر ہ اور پال دوفوں ساتھ سات م ہوتے ہہوں تو پور ےکو جو دیا جاے بیہاں کت کے اس کے دوت م 
موا ہیں اورا کا ایی لت ا ر ےلو و ولال ہوگاء اس ل ےک جو دونل تم مو سے ہیں دہ بای ادرشیرہ ہے اور ای تحت ( کی ) 
ای اددشیرہ ہے بای الما مدکی کے جو مار نے سےشیرہ کے دول تم ہونے کے بعد ای میں انی ڈال گیا ہو ۔ 
اللغاث: 
الکصیر 4 وڈ جو شرہ۔ الخ 4 ا جل دیا - ر ۔ اة بار کرت چا پا 

مک کی شال ے وضاحتف: 

فرمات ہی ںک ال شیر اود پال دوفو ایک سات رشح ہوتے ہوں نو اس سورت میں پان اورشی ‏ ہکایک ساتھ جو دی جاۓ 


ر AN SE ARL SIR O2 Hl‏ 
ادراتا ایا ہا ےکا کا دولل م ہوک ایک لث پاق ر ے جوعلا ل ہو کیرک جود و تلت ت ہو سے ہیں ان میں ی اورشیرہ ووی 
ہیں اور جو ی سے اس می بھی ریثروں میں٤‏ اور جب ایک لت شی رہ علا ل سے بچھر پالی ملا ہہواشیرونذ درج اوی علال ہوگا اور ړا 
مرح ے کے شر رہ اورک ہیا کر دول ت کرو گیا اور ای E‏ اطا گیا مولو ا ہر ےک ووی صلا اور درت 

ہے ایر ماش ہن کی طلا ل ہے جس مس پان ی بھی ملا ہے۔ 


ہے کو واج 5 و 


يا عَقَرَة ارق من عير وَعِشْرَرْنَ دورق من ما قفي وجه الول بطح عتی يقي تسم الجْمْل 
لته ثلث العصيرء رفي الج الماني حَتى يَذْعَب تلم الْجْمْلَة لِم قلا . 
تنک : اس صور تک بیان ے ےک دی پیا شیرہ ہواورٹیں پاد بن تو بی صورت میں پیا ا جاۓ یہا لک ےکک کا نواں 
حص با دو جاۓ ای لیک نی شر ہک مت ہے اور دوسری صو رت ٹیس ( اتا ایا جا ےک )ک لکا دومث م جوا ے ای وک لکی 
وجہ سے جم جیا نکر کے 
مخ ایال ےوضاحت: 

صاحپ بدا ر مات ٠ی‏ ںلقاعدة تاک مال ہے ےک شلا یں رو رٹ رہ ہواورٹیں دورق ای ہو 7 فلت یی نی 
جب نی لے اڑا ہواسے اتا پکایا جات ےک ےکوی قاری نی کا ندال حصہ بای ر ہے ای ل ےکسلیں ٹیس ےلو شر کا مت 
ےہا نواں حصا کا لث ہہوگاء اور دوسرکی صورت یش تی 0 اور شی رہ ات ساتم مو ے ہوں لو ای صورت مل انی 
سب کو اتا ایا جاۓے کے اس کے دو لمت ی ٹیس پیا نے تم ہو جا میس اور ای کلت سق دش پات با راکم ہونے وانے 
ٹیس پیا می بھی پاٹ اورشیرہ دوفوں ر ہیں اور بای دی می بھی دونوں ر ہیں اورحل تکام برق ارر سے ۔ 


N7 2 ہے‎ رو٤‎ 


ت و کو او سے عی ےس ےر سو ا و و س 24 وم تھ 3 ر ا بی 
رالغلي بدَفعَة وَدَفعَاتٍ سَرَآء إا حَصَلِ قبل ان ضير مَحْرّماء وَلوْقَطم عنه النار تی ذهب الٹلغان 
2720003310070 
یَجلء لانه اثر النار . 
لر چہ: ادرایک چرم جو دنا برابر سے جب اکےعمام ہونے سے کے حاصل ہوجاۓ اور اگ راس ےآ کے ی موی 
راس نے جو مار ہا ںک کک دولٹ نشم ہو کے تو عطال سے اس ل ےک یر کا ہے۔ 
وج : 

متلہ ہے س کرش ٤‏ او رکی حعلت کے لیے کے سے اس کے دول کا بہونا ضمرورکی سے اب دومث یک مرج کے 
تم ہوں یا دواو رین مر ٹیس مین تھا ضرو ری ےک ہے پان اور ای کے دول کا تم دنا ای شی رے کے قراو رتام ہو نے سے 
پل ہون پا کیک یہ بات یل یآ گی ےک ہلت اود ت ماع حرمت ا ےلکن راع رمتس ہے :لاگ رحرام ہو نے سے 


چ 


یکل سے پکایا تو مضید ہوک یکن حرام ہونے اورت نے کے بح دای ےکوی فر نیس ہوگا۔ 


A AFL DYED aig 

ولو قطع الخ ا کا مکل ی سک شی رہ کے میس اھکر پکایا ہا پا تھا ین جآاگ یل ری کی کان دوت مم ہو ےکی 

پیل ہگ ای١‏ اب اگر ووشیرہ سے کی اورک ہو آنگ کےەم سے پاتا ہے اور ای کے دول تم ہو تے ہیں ت ا یکا ای ک لٹ 

علال ہوگا کیو جو وول م ہو سے یں اھ( سے لے ہیں اورا یگ او تی زی ے ام لک ری ل تم ہو ہیں 
اس لیے ی لت علال ہوگا- 


د در رە و رط وس ىص وڈ 


وأصل خر أن الَصِيْرَإِدًا طبخ قَذَهَبَ بغضۂ ثم امریق بعضۂ کم تطبخ الب ختی يذهب الثلكان قالسبيل 


فيه أن تاخ تلت الْجَميْع فتضَرِنه في لاقي بعد الْمُنصََ تم تفع على ماقي ب اب اقب 
بالخ قبل ان بصب نه َء ما يعر حباسم قرحلل يانه رة رال عور ہم حتى قب 
رطل تم هرق مِنه َه له أرڪال تاخ تك العَصِبر كله وهو َل ولت وتضربة يما قي بعد المصََ 
وو ر رف تق ر علی تاق ند اقب بالگ ب قل أن بصب ين نَم 
وَذلِك يَسعَة يخر ج لكل جُزْو مِنْ ذلك زان وَتَسَعَان عرقت أن الْحَلال ای ين رطان وَتَسَغانء 
وَعَلٰی ھذا تحرج المَسَایل وله طرق اخرء وَفِیْمَا ایتا به كاي هداي الى تخر عَيْرَقَامِنَ 


و ٤وو‏ 


الال . الله اعلم بالصواب 

زچه : اوردوسرکی اگل ہے ےک جب ش٤‏ او کو پچ ا گیا اورا سکا پچ ح م وکیا برا کا پچ حص ےک راد کی تو ما یک وکنا ایا 
جا ےکا کا دو مو ہے ا کا طریقہ ےس کہ پور ےک لٹ کا لک را سے اس مقدار میں ضرب دیدد وکر نے کے بعد 
گی ہے پھراسے شی ہنی مکردواس مقدار ےت ہونے کے بعد جو بے ےنم موی ہے اس میں سے کا ے بخ لبا ج 
تیمس حافسل ہوگادوعطال ے۔ 

ا کی وضاحت ی ےکر دی ری شی ٤‏ او رکو ای گیا یہا ںج کک ہیک دش نتم ہوا پچ راس میں سے تین ر کر اد گیا تم 
بد سے شیر ہکا نل ےو اور وہ ایک لث او رای تپا ے اور پرا سے اس مق رارش ضرب دے دو جوک نے کے بعد گی سے اوروہ 
مقرار ول ہے انا لی ضر ب ٹیس ہوگا ری ںکوا مقدار شی مکرو ج پکانے سے ہونے کے بعد گی ہے اس میس سے 
کے سے رورا وا ان یت برح کے کے دی ای کے زام نے پان ا شی رو یش سے 
ورور اور رولو ے سے وی علا ے۔ 

٠ اوراس اکل بسا یکی ہوٹی ے اور اک کے لیے دوس را ربت کی سے اور دو ریت نس رکم نے اکنا مکی ہے الع‎ ٠ 
تی کی جائ بکفایت اور ہدابیت ہے۔ وام باصواب‎ E 


7 023 جلر(م) EL‏ رپس[ ہے والی اشیاء کے بیان مل ۹ 


اللغاث: 


اهر یق این راد ینا - ار طال رل کی ے جو ایک اس پان ےکا نام ے۔ 


بی رہ جا ےا باق کا م: 

اس عہارت می تیس ری اک کا بیان س کا حاصل ےسب ےک اکم پکانے سے شی ردکی چو مقدارھتم ہوکی اور ھکر اوی کی تو 
اب ای کی علت کے لیے اس ےکا پا پان پڑےگا؟ت ا سے مم اسل اورطر یت ےک لود ےش ر ہک لت نا لک رکفو اک رلو پھر 
7ئ ےی قات ہوئی ہے ا سے الیک لو ٹکرلو اس کے بعر جومت ا کرای ی سے ا بھی لو فکرلواورگر تے کے بیکش 
مقدار گی ہے ا ےگ یو رکرو ال کے اعد کے اکر سے کے بعد جومقدار بای یکی اس می ا لن تکوضرب روچے لے 
شر سے ال کک اھ جال شرب کوچ دکرنے کے بعد ال قرا ر کردا عم تیم کے ای جس سے 
انی ہی مقداراورجلاکی پا سے تب چاککردوشی رو علال ہوگا_ 

ایک شال یہ ےل ا رر شیرہ اکور ہواور پان سے ایک رل نتم ہوجاۓ مر ہش ۹ر یکر رس 7 
اب بای کی عل کا کی طر یت ہوگا؟ فرماتے ہی ںک اک اصل کے مطابق *ا ررش کا ملت کالہ وتن ۳اک" کال دیا جاۓ اور چھر 
اسے ۴ا ریس ضرب ووتو ھا لی ضرب ۳۰ رہوگ ا ب ال ھا صل ضر بکواس مقدار پٹ مکردو جو پلانے کے بعد اورگرانے کے سے 
پیل تی اور ظا ہر کہ ہی قرا ۹ی اس لیے حاحص ضر ب تن رک۹ ری نی مک ووتو ی صل قے م۹ موک اور مکی مقیرار 
علال مور 

وعلی ہذا الخ فرماتے ہی ںک ہم نے ا بک کفآپ کے سام بیان اور علا کر نے کے کی فا رم نے اورط ری می 
کرد سے ہیں جن ےآ پآسالی کے سا قح سےا لک ینز کر کے ہیں اس لیے تحت ہمز فصل اورسلی کے لیے 
ھا راو رکزلت سی وی وکا مال کی ۔ 


444 


و ابا جلر(م) 7ص .سپ کر اام غا ر کے بیان جن ۹ 


e‏ ۱ ا 6 ہے 


ار 4+ +٭ ہے 


صاحب عا اور صاحب بای ےکا س ےک کاب الاش رہہ او رہاب الصیر دووںل بی ال ط ررح مناسبت کی طرح 
انبا نکوشراب و ی اصصل کول ے ای طرں صید اور شکار بن کی اسے ہآ تا سے اس ان وولو ںکو کے بعر 
دککرے میا نک یا یا ےہر چوک اشر ہیں قرم ت کا چباد نالب ر ہتا سے اس لیے اجقنا بن امع ھی کے پل وکو رنت رر ےکر صاحب 
ماب ن ےکتاب الاش ہراب الصید سے چ یا نکیاے۔ ۱ 

صید ےلو نی :صید لفو ین میں غا رہن وک صید اصطیادمصدر ےن مل ےاور اصطیاد کے 
مت بھی ہیں شک رن ۔ 1 

صید کے اصطلا ی ن : کل ممتنع متوحش طبعاً لایمکن اخذہ آلا بحیلة سحن پروو جاو رجہ طور پرانانوں ٠‏ 
ےڈ ر ہواورحیلہ کے بی اے پل کن ہوا سے اصطلا ج شر میں صی ر کے ہیں۔ ۱ 


د ےر و روٹجھے سر ور رس ور رر و ور و سو ورت تفم ےہ ےر سے 523 
الصید الاصطیاد وَيطلَق عَلى مَایضادء والفعل مباح لغير المحرم في غير الحرم لِقَوله تعالی #إوإذا حللتم 
رست رور د رودو ٹرد روووو وومع 


فاصطادوا4 (سورة مائدة : ۹۲) وَلِقَوَله عَرَوَجَل وحرھ علیکم صیں البحر مادمتر حرما (سورة مائدہ : )٩٦‏ 


O04‏ 3 کے سد -- رهه سای ہے ےےل ا اور 2 س 3ے 0 رو س د 
وقوله عليه السلام لِعدی بن حاتي ا ئي چ اذا ارسّلك كلبَك المعَلم وذكرت اسم الله عليه فكلء 


ےد کات دو ر بے د ٤‏ و ت بے ےوڈش۔ 


ر گوےر ہے ۔ 7 2 ےت ےت ر3 ٍ ار 
وَانْ اگل من قلا تاکلء انه تما امس على فیهء وَإِنْ شَارَكَ گك کلب انحر قلا تاکل قانك اِنما 
ہ ا5ے سا ہس رووا کے تا ص١‏ ے۰2 سے ^ ہرس ا مر رسای و وت کک و ا 
سمیت على 2 كلبك ولم تسم على کلب غيرك» وعلى اباحته انعفد الإجتماع» ولانه نوع ا ساب 


ا 


مر م 0 80+ 4ص 771 ا 2 CF‏ س 7 کس س ا ہے گے اہ 
انتفا ع بما هو لق للك وفيه استبقاء المکلف وتمکە ا اقَامَة التکالیٔف فَكانَ مَباگا ب ہمز لَهُ 
ر ی لد زی َ‫ ۳ ر ارک ۴ سے سے ل ا ت 


ر ابا یں چھ رج جج رعسعاص 
وکاب من خرن تب لان اعت فی اش رارح لی في لوط لري . 
تنجد: سیر ےکن ہیں شکارکراءاو ھی شکار کے ہوے اور پر ا ںکااطلا تی ہوا ہے اور شک کرنا نرم کے ےن عم یش 
اح ہے اس ل ےک ارشاوغداوتری سے جب تم علا ل ہو ہا تو شکارکرو'ادرابقد کک کے ال قربا نکی وج سے” ج بت کت لوگ 
اترام میش رہواس و تک تم یک شگارکرن ترام ہے او خضرت عدری بن حاتم طا لا ےآ ون کے ای ر ا نکی وو ےک 
جب تم نے اپنے سدھاۓ ہو کک وکو اورا پر ال کا نام لیا فو ا ےکھاؤ کان اگ رشکارمیس سے چ ےکا کھا ےا م کاو 
کیوکمہال نے اس شکارکو اپنے لیے روک لیا ہے او راگ رتمہارے کت کے ات دوس الما ش ربیک ہو جا نے فو بھی د ہکھاہ انس لی ہکم 
نے اپنے کت پرحیہ پڑھاہے اور اپنے علادہ کے کے تی کس بڑھا ےء اور شکارکی ابا حت باھار ( بھی ) منحقد ہو چکا سے اور 
ای ل ےک یراس انود س ےکھانے اداع اھا ےکی ای کم سے جے اللہ نے اتا کے لیے ید کیا ے اور ای میں مکل کو بای 
رکھنا اورا سے ملیف ان مرن ےکی ترت د ینا( بھی ) ہے اذا این مک ےکی ط رح بھی میا موک ۔ 

رووا امھ جن پت تل ے لی یں: 

(ا) ن بی سے ایک جار سے کار کے بیان ٹل ے۔ 

(r)‏ دوس کی تیر سے شکا ر کے جیان یش ے۔ 


الل 


رسال ای کت یبا لغار یھ وڈ ۲ مسك ) روک نے۔دلاسضی تسمی ےی نام لین نام رکا کک اللہ بڑھنا۔ 


6ٌ 


0 اخرجہ کی کات الصید حدیث رقم: ۳. 
شا رک ت ریف اورا سک شی یت : 

صورت متلہ ہے س کسید کے دون ہیں (۱) کا رر ( ۳ )خا رکیا ہوا جانورہ اوش٦ل‏ صی رعلا ل اور پان ے الہ رم کے 
ےکی کی اورخی ررم کے کرم کے اندر کا کرت چا یں سے یوگ رآ نکم نے صا ف طور رای ےکر دیا سے چاچ 
ارشاد ے ”و إذا حللعم فاصطادوا“ جب تم اترام سے لال ہوچاؤ ت شکارکر کے ہو معلوم ہو کرم کے لے فشک کنا مغو ۔ 
اور ترام ےء دوسری چ فر ایا گیا ”و حرم علیکم صید البر مادمتم حرما“ من ارا مکی حالت ٹیل محرموں ےی 
شکارترام ے: شکارکی اباحت پہ ہے صد ہش کی دل ےکہ ج تاب می کور ہے اور می ںآ يف نے صرت ع کی بن مام 
طا لپن کو ہہ ہریت فرمائی ‏ ےک اکر کم ادڈد پک اس کک وچو تے ہہواو رکا شکاررجس سے پک کھا تا سا دہ شکا ہا رے 
لال ےاوراس مل ےک کھا کے ہواوراگر خا رکردد چاو رش سے پک ےک اکھا لیا ہے باتہارے کے کے اتی دو اکا بھی 
اس خکار یں ن رک کرجا ےل کان ےکی اجاز یل ہے ءا حد ہت ںی لفط ”فک“ سے فا رکی حلتدداباحت ونی ے۔ 
وعلی اباحعہ الخ فرماتے ہی ںک شکارکی اباحت پر اص ت کا صاع بھی مضعق ہو کا ے ادر ابا شرعیہ یش سے ایک 


0 ہے بلر) EOE PIR‏ امام غار کے مان ی . 
توئ جت ہے شس سے علت وترم ت کا شمدت ہوسا ہے۔ ۱ 

ولأنه الخ شےکارکی اباحت شی وکل ہے س ےک جانورو ںکوانْسا نو ںکی منفحعت کے لیے پیراکی ا گیا ے اب بے ضفعت انا 
سو شر ہا ود یلت ے اور 

سے میالیف یں مکلغات کے تم کر نے بقرت دبا بھی سے »کوت اکر ملف اگ لکواضیا می د ےگا اور چا لور لاک ہ کر 

سو پچ رانما یکا ات وا ادا کا کے کردم ہو جات ےگا اس یچ اس جوانے ےکی فار 
کر چامزاورمیاعٗے۔ 

ٹم جملة الخ فرباتے ہی کا لک ناب کےتمام احم وس ای دوفصلوں پتل ہیں جن میں سے یی ل جوارع ن 
شکارکی جافور سے شکارکرنے کے بیان ٹس سے اور ووسر ی صل رووا سے شکار کے بیان مس ہے۔ ج انشام ای ارت بآپ 
کے ساس ےآ رہاے۔ 


OO 


ر SES O2 i‏ سج جججر ءےعرہر 


فَضْلٌف الْمَُوارح 


کل ششکاری جانوروں کے بیان میس سے 


ھی چت رسعو لآ پ نے بڑھا ےک اتاب الصید میں ووصلییں ہیں: 
#۴ فصل فى الجوارح 
تان ون شش بے ی اوا مان ر ن ار ی پر مقد مک ےکی وج ہے ےک 
جوارح یوان ہوتے ہیں اود ری جماد ہوناے اورتیوان نے ای ے اس لے مان 8 یں اش ےا 
اتضلی تکو ہائی اور برقرار رک اگیا ے۔ 
ور ےک ہجار بار کی ع سے جس ےن میں کرنے وا 


3 


رو تی ڈٹ ٹر مت 7 الضَفیرِ رَکل 
ITF 7‏ کی کے ا ا 2 7 ڈو 
شىء علمته من ذي ناب اليسباع وذي مخلب من أ زر اباس یضَیْدہء ولخي فما وی ذلك إلا أن 


ذر2 گات وَالَصْل فيه وله تعالی ظط المع من لوار مگليین) وَالْجَوَارحٌ الكرَاسِبٌ في تايل 
دو رر 


المكلبين المُسْلَطِیْنَ قیتتاوَل الكل بعمرمه کل عليه مَارَوَيتا ِن َيب عڍي اڑا » وَاِسُم الگلبِ في 
لتو قعل کر سی ئی تی وای نت ا تی بن انه فلت ان 


اک ا 


لايعملان لغيرهماء الس لعلو ھی لت لخسامیه؛ وَلْحَقَ بھما ب بَعْضْهُمْ الح ب0 لہساستة؛ 


O E‏ لن انوا من النتض 


صپض ہے* 


ينطق باشْيرَاط التعلیْم > وَالْحَدِيْبِ به بالرْمَالء ر اما صر اله بالتغلیٔم لیَكُوْنَ عَايلًا له فرشل 
بازساله ومک عَليه. 


زچه: فرماتے ہی ںیک سد ھا ٢ے‏ کے ےہ کی سے باز سے اورتمام سکھاۓ ہوئے زک لکھرنے وائے چانوروں سے 


7 نا جلرزم) EEA DIOR‏ اام تکار کے یان س ( 
کا کنا چا تا ہہ جا ع صنی ریس س کہ ہردہ جا ور تم نے سکھا دیا خواد وو درنروں یش سے داخت والا ہو یا برندوں یں پچ دالا 
اس سے غا دک نے می ںکوئی مر ٹنیس ہے ادرا کے علادہ می سکوئی تریس ہے الا یکم اس کے ذ کو پل اورا سلس میں اللہ 
مال یکا یف مان گل ے ”وماعلمتم من الجوارح مکلبین“ اورا تول طا جوار خکواسب (عمائ یکر نے وانے ) 
کے مع مس ے اور مکلبین مسلطین کے میں ہے اہنذابیفر مان اہ موم کی وج سے ہر جار ںکوشائل ہوگا اور اک موم پر 
0- 900 لوق چ اوراز رو سے لفت لطاب چردرندہ پر وا ہے یہ یک کک 
شر گی 
نام الو لوست واو سے مرو س ےک اکھوں نے ا موم سے شیر اور رہ ھکا اسشا کیا ہے »یوک ہے دووں دوسرے کے لیے 
کا می ںکر تے :شی را؟ فی ئک یکیو ا نک کون ٭او رح مات نے شی راور یھ کے س تھے جقی لکوگٹھی ملا دیا 
ا 7ص-صص ی ا »ا لی ےک دوخ س ان ہےلہنرااس سے اظفاغ ہا یں ےہ : 
پھر( انورو ںکو) سکھانا ضرورکی سے ال لی کہ جوا تلاو کرو وت صلم ےط ہے بر ولال کر گت ب پک (ماری 
زا س م ارال رولٰوں کے شرط ہو نے پردلاا تکرری ے٤‏ اوران لک یک قاری جانورسکھمانے سے بی 
کہ سیر وکا ا کہ وہب کک کے لیے عائل بے اور ای کے چھوڑ نے سے دوڑ پڑے اور شک رکوا ی کے لیے روک سے ۔ 
اللاث: 
بلا دامت۔ لبا ع درنرے پر ھا ڈگ نے وا غئے۔ 7+03۸ رالاس4 شر 
الدب رھ ۔ ساس کش بن ینگکی_ 
جاندروں کے ر لیے شا رک رن ےکا ۰ 
صور تی متلہ ہے س ےک جوارح اور ز کنن و جانوروں سے شا رکرنا چائز اودمباح سے واو و وکا ہو ی چیا مو باباز یرہ ہو 
اہ ے جانورسدھاۓ اورسکھاۓ ہو ۓ ہوں اورتہیے پڑ یکر میں شکار کے لے بچھوڈ گیا ہونو ا نکا شک رعلا ل سے٢‏ اما مھ وٹ نے 
امام تہ وری وی کے رز سے ہہ فک جا مع ر گرم اختیارفرماتے ہو کا سے یز والا چاّورخواہ وه دررول شی 
ے ۶ ا نول ت ا ا واگ ےل ال سے شکا رکرنا علال اور مہاب سے مین اگ ان ہی ستعلیعم یہ ہواورآھھیں 
سمدھایاجھی گیا مولو پچ را کا کیا ہوا کا ر ملا لکل ہے ہاں اران ےغار کے بعد چانو رڈ ندم د پا اورکی انیا نکو لگا و فع 
کے کے بعدووعطال موک کر بروان فع علا لی ہوگا۔ ۱ 
والاصل فيه الخ فرماتے ہہ سک شکارکنندہ چاو رو ںکا داشت اور پچ والا ہونا اورا کان لیم اف ہونا ورال ر آنکری مکی 
ال آیت سے روط سے ورگ آیت ال طرت ے ”یسئلونك ماذا أحل لھم قل حل لکم الطیبات وماعلمتم من, 
الجوارح مکلبین تعلمونھن مما علمکم الله فکلوا مما أمسکن عليکم واذ کروا اسم اللہ علیہ“ ن اے ی لک 
سر ار کے ہی ںکہان کے ےکی چ زعلال ے؟ تو آپ ف ماد س کہا ر ے ے اه چزو ںکوعطا لک یا گیا ے اور جوم 


7 آنْا بی جلر(م) ان ےا AE‏ اکم ہشکر کے بان بش ۹ 
ھا شکارکی جانورو ںکواس حال می ک وہ مسلط کے کے ہوں (شکار پر )تم ای سکھا اورا پر ای کا نا لوہ ای آم یکر یی شوہ 
ارگ ب ںآ گئی ہیسں جو غا رک اباحت اور ا سکی عات سے تلق ہیں کیو ہق رآ ن کرم ے احل لکم الطیبات ر وماعلمتم 
الخ کا عط فکیاے او آم کر یکا ہوم ہے س کہ ا یں بھی علال ہیں اورسدجاۓ ہوۓ چاورو ںا فک ری ال 
ہے اور پھر لٹا جوار مکواب ےمم جس ( ما یکرنے وانے) سے او میں مسلطین ےن میس ے لپا اس سی کے اعتبار 
71 یت عام ہوگی اور ای میں پروہ اتو رشا ٣ی‏ اور داشل ہوگا پتوہرھایا ہواہ+واورا سے شکار بر مسلط اکیاگیا بو اورا گم کرت 
غرل بن ا کی E‏ رال گرری ے کوک انس یس لف کک بآیا سے اوراشت مل ہردرنرے کل بک اطلای ہوا سے 
ہا ل ت کشر پک یکل بک اطلاق ہوتا ے چنا خی بن کے حل قول ےکم ہآپ نے جن الواہ بکو بردعا دی ہے 
رای تھا 'اللھم سلط عليہ کلبا من کلابك فسلط عليہ الاسد فقتل“ کی اے اننا بد نت پر اپےکلاب می سے کی 
کل بکو مسلط فر ماد سے چنا چ ایند نے ای بر شی رو مسلط فر مایا تھا اور ای نے ا ےم کروی تھا اس سے معلوم مواکے ہرد رن وآ یت کے 
موم میس شائل ے او راگ ووسدھای ہواہ وذ ا یکا شکارعطال او رمیا ے- 
وعن ابی یوسف بای الخ ا کا حا کل ہہ سکام الو لوف واشمووماعلمشم الخ کےموم سے شاور ریک اسشا 
کرت ہیں اوران کے ڈر یج شکارکرن ےکوعطا ل نہیں یکت کیو شی بلند ست موت ے اوک یکو ناطرس یں لاتا ج بک رچ کین 
اورشں ہوح ہے چناغچہ بے دوو ںای دوسرے کے لی ےکا کیو ںکرتے ء اذا ان سے شا کرانا مل ےش لوگویں ے 
ضرابت اورینیکوعا ارذ ےک رگد ادر لک آعم یک لکوم تن کیا ہے۔ 
۱ والخنزیر الخ فرماتے ہی ںک ف زیا سب کے یہاں سی ے اور رت ات ان ا ا 
کک بھی جوائے سے اس سے اٹھنا ہا میں س کیرک اتا ا اس مرامے۔ 
۱ ثم لابد الخ ایکا ماگل ىہ س کردرندوں اور پرندول کے شکارکی علت کے لیے ا ن کالم یاف اور شکار برمسل کیا ہوا 
وا شرط اورضرورکی ہے اس لیکن ق ۲ 1 وماعلمتم من الجوارح الخ اورحریث إذا أرسلت كلبك المعلم کی 
اورارسال وولوں چ ری مات میں اذا بات صید کے لیے بیدونوں چ رر ون ات تروک ہہونے E‏ 02 
ےکم کے ھال رآلے ضار ۓگا اور زی دوانسان ےق مقام ہوا ےگ اور ا کے یلیم یاف مون اورا ورذ 
سے داقف ہون ش رما ہےاپذا اس کے قائم مقام ی ہا ور کے بھی یم بات ہوا شرط ہوگاہ کہ وہ انا نکی ٹاہ کر کے اورا 
ےار ےی جاور پیٹٹ بپڑےاورا ےکچ کہا سے ما تک اورم۳ع۱م کے قرموں می چھاورکردے۔ 


م روو 3 وراو 2 سا ےا ت 2 3س 2ے و 2 یں ا 
ال وتعلیم ا ان يرك ا الكل تلاك مَرَابٍء وَتعلیم لازي أن يرجم وَيْجِيْبَ اذا دعوته وهو مائو 

د س الله ء اپ مو ا و 3 سب ء3 ا اث 2ے کے ك 
عن اہن عباش چچ ول بدن البازي لايحتمل الضرْبَ ب وَبَدَنْ الگلب يَحْتمله فیضرب ليتر که و نة 
و و لے ور ر ر ر وی کے )ي ری 9 ومسو 7۸7 ڈو وروي ۱ 
مو وت عادة» والبازي متوجخش متفر فگاتتِ الإ کا نيه آما لکلب هر لوئ 


می1 4 


مالوفه وهر ال کل وَالسْيِلابُ. 


و لے ©_ 9 r‏ اکا م غار کے جا نکی 
زچه: را سے ہی ںکہ کے کی م یی س کہ دہ ن مرج کھانا چو د ے۔ اور با زی م ہے ےک وہ لوٹ چائۓ اور جب تم ا نے 
بلا اوہ جواب دے اور رت ابن عپاس وائ سے منقول سے اور اس سل ےک کہ با زکا بدن ٹاک ی کا ابا میس رکا اور کے کا 
بدن ضر بکا اال رکا ہےء ہنا کو بارا جات گا اک و ہکان کچھوڑ د ے اور اس لی ےک شی مکی علاصت اس چ کو کک نا ے جو 
ا لکی عادت رتوب ے اور پاز (ازسانع سے )موش اور شر موتا ے اپا ا یکا جوا ب د ینا ای کے کک جا ےکی علاصت وی ریا 
کل ب نو وہ عادحا لوف ہوتا لپا ای کے کک کی علا مت ا کی مرکو ب چک وھوڑ ن ہوک اورو وکیا اور اچنا ے _ 

اللغاث: 

مالو ف ) مانیں عادت اور مول وخیرہ۔ مر خش 4 بر کے والا اور انُالّْوں سے ووررۓ والا_ الإ جابة ن 
جواب د ینا کی جات کو مان لین اورک برا ہوا ۔ ڈڈالا ستلاب چا چن ٭اٹھاتا اء ینتا 


ٹکار چانوروں 7 ام کی صورت: 

مورت ستل ہے س ےک شا رک نے دانے جانورو ںکیاعلی مک یکیاصورت ہوگی؟ تو اس لیے میں عو مہ ےک ہ کت اور بازی 
م اورطر رتم مس فرقی ہے چنا کے کم تو اس ط ر جوک کہ اسے اتا مارا چا ۓےکہدہاپناشکاکردہ اتور و0 
کم تن مر ای سے پیل صاد ر موی تن مرج دہ شکا روپ کر چھوڑ ےلو ےکی EE‏ اف موی ہے را اسے شکار 
کر ےکی ست داورسار یقلت دیدگی چا ےکی ء اور ہا کی کی کا طر لہ ہے س کاس ےا تا مایا اور س ایا چا ۓےکہ جب وہ ا ڑگر والیس 
ہا ےو بلانے ہلوٹ آ کے ار باز یں رضت باہو جا ےا ا ےکی م اف رار د ےکر کا رو تھی ےل ادب 
تاب فرباتے ہی کا مک بیط یق راودا کی ورت رت این عا سے کی مرک سچ اورم و فرماتے ہیں وبه نأخد 
زفرقرل آی فة اید (نااا/٢ء٥)‏ ۱ 

ولأن بدن الخ ا کک ای رن ی اک وو ےک کت مارادر غا یکو برداش تک رسلا ے اور 
ا ےتھک شا کرای کم د ینا آسا نا اور نا ےا سلا کےان میں ترک اک ںوکلم شا کی گے ا 
کو پرداش تاک رکا اپ زا ای کے تن می صرف پل ٹ٦‏ ےکوی تم شا رکیاجات ےگا ء او ربچ یہاں مکی علا مت ہیر ےک جا پور 
ابی فط ری حادت سے با زآجاۓ اورم کے اش سے وہای مرقوب اور نہ یہ چ رکو ےک کفکردےء اب کے کی فط ری عادت چوک 
ا یکا شکارلوکھان اد راوتا اورا کنا ے٢ل‏ اجب وہ تین مرچ شکا رک نکھاۓ اورا کی طرف نہ تو ی کچھا جات ےک کرای نے انی 
فطرت برل کی ہے اورک کا ای ےکہرا ا ہڈا ےءاسل لیے کتے کےیتن مس عرم اکل اس ےکم یافت ہو ےکی علاصت بوکی ر ا 
ستل با کا اؤ وو فط رت ازمانوں سے حخظراور مو ہوتا ے اور انا نکی شکل تو وور کی بات سے دہ اسان کے سا سی بی سے 
کن کرو ا انا سے افوں ہوجاے اوراس پانے پر جا وی ھا جا ے٤‏ کک م یاف وکیا ے ادرا را سے 
قائل ہو چک کر 


ر ظر لاس رػ را ے <5 ر ٭ھجج اللو ث بب يثٹثر ‏ ۶ی 


م رط ترك الل کان وها عِنمَما وهو راي عَن آبیٰ حَبْفة اا لن فيما دونه مَريْد الإحَیتَالِ 


و انال جلر(م) RSENS‏ ام غار کے بیان س ۲ 


سے می را ےھ ا سے کو 5ء5 7 ہے ر سے سر ا اک ra‏ ت Gd‏ 5+ 7 و3 و 


فلعله ترك مرة او مرتینِ شبعاء > دا ترگ تنا َل على ته صَارَ عَادة لهء وَهْذَا_نٌ الثلات مَدة طرِبَبُ 


للاخیتار وابلاءِ الأَعْدًار گما في مَدَة ايار رفي بعْض قصص الخيار» ون الكثير هُو الذي يع مارة 
على الم ُن اء وَالْجَمْع هر اكير راذن الت بء عند أبن ييف ا على مادگر 
في الصلِ يبت 2 ت العليم مالم تعب على طن الصائد انه مُعَلّم يقير بالات .قيلعت 


ہیس ہے 9 272 >پ ور ٤و‏ 


اا اا ا کی اتال کنا هر صله في جنسهًا. 
۱ تنجد: رایام تہ دریی ول نے تین مرج بچھوڑ ےکی شر کا ہے اور حرا ت صا یں کے یہاں ہے اور می امام الوصیف 
لٹ سے ایک روات ہے یرگ اس س ےکم میں مز یړ اال ہیں اور ہوسکما ‏ ےکم یر موس ےکا وچ سے اس نے ایک پا دہ مرج 
بچھوڑدیا ہو لن جب اس نے تین م بجھوڑ دی تو ا اع کی وکل ہوکیا ککھوڑنا ا یکی عات بن کی ے اور یراس وج سے سے 
کات اک ت ہے جےآز مان کے لے اوراعذارکی جا کے لیے مقر رکیا گیا ے جیے مرت خیار اون اخیار کے واقعات 
ال فور ےن 

اوراں لیے رکش ری دومقدار ہے جع مکی علامت ہک سے نہک مل اورک جع ہے ج٘ سکی ادف مقت رای چپ ماو 
ٹین کے متمق رکیا گیا ہے او سوط بیس بیا کرد ورا حت کے معطا بن امام اب حلیقہ 2 ھی کے یہاں اس وق ت تک لیم اب ت یں 
موی ج بک عا ری کےکمان ب می ال بیس ہوگا کہ وکلم اف ہوگیاء اس لی ےک مق دمہاجتتباد ےکی پاش اور ماع سے 
معلوم بون ہیں اور ہا کو ہا یں ہے اذا ا ےکی بدا بمو دیا جات ےگا جعی اہ اس رع کے مسائل میس امام انم 


طضبع پا سیر ہوناء پیٹ کر جاا۔ فطضربَت پچ ےک یگئی مقر رک یگئی۔ الا حبار ۲ز اش اتان جار برکہ۔ 
طڑالمقادیر قدا ر یں مقر ر کے ہو ے أمور اتفویض پچ رہن ونیا ا 
شکاری جانو رکم کے ایی اصو لکا بی متظر: 
فرماتے ہی ںکہ کے ےم اف ہو نے کے لیے اکا ی مرجب نہکھانا جو کور سے وہ درقیقت رات صا ن کا ملاک 
ہے اورامام پأفمم زط کی الیک رواییت سے اورا ںکی وکل ہے ےک تین مرخ کم ٹس یراتا ل سک وکا ہ ےک کی اور نز سے 
یہو ےکی دج سے ایک دوم رجہ کے نے شکارچوڑد یا ہوا ن اگ تین مرج ای نے ای کیا اورا کو زکھای و اب ھا جاۓ ٠‏ 
کک وم اف ہوگیا ہے اور شک رکو نرکھانا ا کی فط رت بن بی سےء او تین مرکو شرق ارد بی ےکا دچ ہے س ےک شلا ت اسک مت 
ے کے شر لت می لکئی مقامات بآ ز مان اور ہا دغیبرہ کے لے سی کیا گیا ہہ چنا یہ صاحب وناب ےکسا ےک حطر ت موی 
وخر ا کے وا تے بی ںبھی تی ری مرح رحفرت موی علیہ السلام ن ےکہا تاک إن سالعکث عن شی الخ ای رح شرلیعت مل 


7 آنْا با جرچج EASE SIOR‏ اکا شا رک مشش مم 
مت خیارشین دن ے؛اقلش رست مش ین دن ہےء تمتعوا فی دار کم ثلاث ام ںی می نکی ھت ہے۔(تایا/ ۴2۸) ای 
مورت تلہم فی مکی چان رشن کے لے بھی جا کو مدت مق ردکردیاگیا۔ 

ولان الكغير الخ E‏ ای تی نک ےکی دوس ری وسل بر کم اد رسکی کی علامت ش کی رہوکی نہ جن 
کو غلا ماوت کی کا نموت اورصدور ہوسا سےء اس ےکر یکول مکی لام مقر رک ر یں کے اورک رمع ےیک اوی 
مقدرارہحلاث ہے لزا شلا ث دفو < کوک اورم افد و ےکی عطاصت اور وکل قرارد یں گے۔ 

ا 82 سج کت 

فرات امن بے کاجقول ے وی دا کم و ا ایک ردایت ہے یہاں ی تار چ ہی کراس سللے یں لام م ید 
SS‏ بے غاا بآ جائے کا تیم اق کیا2 ' 
وم یاف ہوگاور نیس ٠‏ اور ا کو ماد پر وو فک کیا جا ےگ اور جب اے اتا لی ما قین پان الب ہوگا اس ونت کے 
م اق راد د ےکر اسے شیا رک ےکی رارکت اور انار ٹی دید ہی گے اوراس طرح کے اکل میں امام ام وٹ کا نی 
ضا کو ہا ےی ہہک رائے وڈ ر ےے یں ۔ 


وَعَلى الرواية ة الى عِندۂ (أبي خَييْقَة يماي ) يحل ما اصا2 هالت رَعَنْتمَمَا لاَحلٌء اش 
سے اللاب وليل سے ہپ ية كلس ےا و رش 
می 


فی سُکرّتِ الول ء وله أنه اة تعْلیْمه عندَه گان هذا صَيْدَ جا رحو مُعلَموْ بعلافِ یَلكَ الْمَسْتَلةه ان 


ر کت و 


ادن اغلامء » ولا يَحفق دون علم العَبد وذلك بعد المباشرة. ٠‏ 

تنجد ذ اور یکی رواییت کے مطابق امام م وی کے بیہاں وہ شکارعلائی ے جو کے نے یسرک دق کیا سے اور صا مین می ا 
کے بیہاں علا ل یں سے یلا یل ہونے کے بع ہک تیم یات موک او تیم سے پیل دوقو نیم یاف رےگاءل پا یسر جائل 
کت کاشکار ہوگا اور ہراس تصر فک طرحع ہ وکیا جومول یکی نا موی کے وق کیا پا ے حط رت امام انم ولیہ کی وکل ہے س ےک یری 
رہہ تکار کے وشت رکھانا کے ےم یاف ہو ےکی علامت ہے اپ تیسراشکارسدھاۓے ہو سے چاو رکا کار ہوک برضلا ف ا سے ۔ 

کے ا ےک اطا چ ادر اطا لام کے ہا سے انی بد اا رک لئ بارت کے بعد چ 

اللغات: 
ات صطاد4إب افتعال سے ا یکا عحیضہ سے طا ۶ےہ بل شدہ ےکن : شک را ال مار چ باو را ست 
کا مکر ے والا۔ 


تیر ونوک م کا حص ہے یلم یکا مکا؟ 
ورت مہ یہ ےک امام اشنم ول کی وو روات جوت را ت صا سو اط رح جاک جیا کاب کے سے 


ایا 2۱ء AFL ESL‏ رصع اض ے۲ 
تن مرحبہا کا شکار نکھانا شرط ہے اس روایت کے مطا بی یس ری مرح کا چا ہوا شک راما ا کم کے ییہاں لال ہے جک 
ضرا ت صا دن با کا لک ىہ ےک تن مرچ کر زہکھوانے کے بحد چوک مرخب کا شکارعلال ہوگا ان حرا تک وکل ہے ہے 
کہکتا شن متیر کا رک کے نکھانے کے بعد دی ام او ریم با شار ہوا ہے اون مر عدم اکل سے پیل وہ خی لم ہوا ہے 
زا تیسری مر میس ا کا شکا رک چنا کاب چان ل او رکاپ خیرم کے ھا رک ےکی طرحع سے او رکب خی رمعل مکا کار حلا لیس 
ہے اپ کلپ محا کا تیسرا شک رجھی ملا کیل ہوگاء او اس ER A EL‏ کا 
وہ نامو ران مول ی کی ہے خا گی اس تصرف کمن میس اجاز یں ہوک ہلآ جرم کے لیے اچاز ت موی اور غلا مکا تخرف 
گی اورواجب الردہوگاء اک طرں صو رس سیل میں کی کت کا مسر اکا رعلا ل یں ہوگا باک جب تس ری مرح عدم اکل چا گال 
آَیرووالا شکارعطال ہوگا- 
وله الخ فرت اما نشم ی کی یل ىہ ہےکہ جب کے نے تیم ری مہ کا ڑا اور سے ہایس ایا تو اب ا یکی 
طرف سے من مر عد ماک لکاتقن وکیا او رن مرح کھانا ی صلی صی رک شرط ےلپ اا کیا تی مرج شارکرن اکپ عم سے 
شکارک رن ےکی رح ے اورکلپ مع مک شک رعلال سے لا سک کا رشا رک علال ہوگا۔ 
را دو ملس سے صا کی ٹا نے اتشہا دکیا ہے نو ا کا ال کے سے اتتشباد درس تکل ےکیوکہاذن نام سے 
اطلاع د ہے اد رآ گا کر ےکا اور جن بتک مہا سے وا کو یا ال کے یس ملا مکو ازن کی الا میس ہوا اس وق ت تک رذن 
مکی ہوک او فلا مرکو ییا طلا کور تقرف کے بعد موی لا ا یکا تصرف جوااس نے مو یکی نما موی کے وق تکیا ے مور 
گن انتقصر فک تصرف ے او رکو رگن القر فک تصرف ناف زکہیں ہوتا اں لھ اس نےگرصورت مل قا کر درس یں 
(nelle)‏ 


کر وور س 


شش شش شس سش شش ر 
َال وَادًا اسل كله المُعلم او بازیة وذ کر گر اسم الله تَعَالی عنة اِرْسَالہ فَأَحَدٌ الصَيْدَ وَجَرَحَه قَمَاتَ حل 
و 


سر3“ 1 E‏ 
َ َو من - حَدِيْيٍ دی کک ہی 


رچه:زے ہی و مت کے ونت ال کا نام لیا 
چنا جاک نے خا رک رچ زک اسے نظ یکردیا کر شکار گیا فو ا سکاکھانا علالی سے :٦رت‏ ع دک جن مات کی عد کی وجہ سے جم 
دوا تکر گے ء اورا لی ک تایا با زرآلہ سے اور استعالی کے بغی رن آلہ ے ع الت ہوگا اوران دونوں یں استعال ارال 
سے موک لپ اا رسا لک وج کے او رر چلا نے کے در ہج یش اتا لیا ہا ےگا اس ےا رمال کے کے رور ی ہے۔ 

اور اکر جو لک ری نے تمہ چوڑ وی تو بھی علال سے ایی کے ماب جم یا نک کے ہیں اور جان بو چ ےکر تم 


و نال جلرنم) 27 SACL‏ اکم ار کے بان میں ( 


چو ڑ ےکی حم تک وکا ب ال انیس ییا نک کے ہیں- 
اللات : 


کلب کت فإبازی) بان کرہ۔ لی پہ ترجیکنا۔ رار 4 چلا نہ کرا۔ لال کین ری پات 
ل[الدسمية )م اش ڑھنا_ 
غکاری جانو رچھوڑے وت مم ال کاٹ ے: 

مورت ستل ہے س کہ جب غار نے اپنے سدجاے ہہوئۓ کے ا با ڈوم با کر کار کیا اور ای نے ششکا رک چ کر 
ا سے یکردیا پچ شکارم مکی تو ا لک اکھانا لال ے اور ہا ت ے > کیوک خضرت ع ری بن جام کی حد یٹ مل صا ف طور پ یضراحت 
ے إذا أرسلت کلبك المعلم وذکر اسم الله علیہ فگل۔ 

اس سمل ےکی ی ول ہے س ےک تس طرئ تیراو رکچ ریذن کا آلہ ہیں ئن چلا ۓ تما ے اور استتمال کے خی ران سے ذر٤‏ 
مال یں ہوتا ای طرح شکارکی جا در ضلا کا اور با زی آل زی ہیں ہلیان پرون استعال ان سے وج نف میس ہوگا اور ا ن کا 
ا تھا ل ا چھوڑنا سے اک ل م ہے ےک ہاگ یں چو ے وق تی پر کی ےا برا نکا شک رکیا ہا او رعطال اورمباح 
ا(استمال ے۔ 

ولو نر کہ الخ فرماتے ہی ںک اہ بوق ارسال شکارگی ے توت ہوگیا تو ا یکی دو عاس ہیں )١(‏ غ اوت ہوا ہے 
(۴) یا اسیا ہوا اکر یہی حالت ہومیی ع رآ تم ےت ہوا ہونذ شکارترام او راگ ناس چو گیا موتو شکارعلالی ہے جیی اک کاب 
ال ہا سا سک فی ل1ہی ے۔ 

و‌ “اڈ 7 بج ار ےه رھ ?ووو دیس و ۸ و 

نے س يي گام الرواية ليت رک وت اي زع کان ون ادن 
باساب مَاوُجد مِنَ ایال اليه بِالاسْعمَا سُعمَالء 7ت اهر وله تعالی ظ وَمَا با علمتم من الْجوارج4 (مسورة المائدة:٤)‏ 
ابعر الى شراط اجرح ذا هي الْجَرُج بمَعْتى الْجَرَاحَة في تايل فَیْحْمَلَ عَلی الْجَارح الاب 
بتابه وَمِخْلبہ؛ وتتافي فى الَْمعء وفيه اخ باليقين وَعَن آي يُوْسُفَ ت ا انه يشرط رُجُوْعًا إلی 
التاوبل الاوّل» وَجَوَابَه ماقلتا . 
رچه: ادا ہرالروایہ کے مطالقی نگ یکرنا ضروری ےتک ذکات ات ای ی وا ادو ع خاد یدن ےکی 
صے میں ہو ااں لی کہ ج آل موجود ے وو استعال کے ڈیہ خکاری کی طرف وب ےء اورثر مان پارگی وماعلمتم من 
الجوارح کے ظا رش دہ نز سے جوز یک ےکی شر کی طرف شیر ےکرک جرح ے تن ے جو ایک تاویل یس جراحت 
ےی میس ےلپ زا ای جار پو کیا جات ےگا جو اپنے دانت اوران بن ےکا یکر نے والا ے اور دوفو ںکو یش کے یل 


ر ابس یہس چججوجر ےنب 
کو منافا ت یں ہے اور اس میس لنقین پر لکرنا ہے٠‏ امام ابدپیف ولا سے مرو س ےک ز یکرم شر !نیس ہے مکی جا وی کی 
رف رج کر ے ہے اورا یکا جواب دای ہے جو کم وا نکر ہے ہیں- 
اللََاٹ: 

لر لجر ز یکرناء کاغاء خون ان - دة و ۔ طاتاب اط داخت۔ المخلب ) پچ 
پرنرے وی رہ کا۔ 
شا رکا زی ہونا رو ری ے: 

صورت مسل ہے س ےک شا رکی علت کے لیے اہ رار وایے کے مطاب کلب اپا زک کا رک زگ یکرم شرط اورضروری سے یوک 
علت صید کے ےڈ شرط ےخواہ ووی ہو ی ون اضطراری ہواور تکار س وع تأقیککنکنیں ہے اس لے زع اط رار ی ے 
کم لیا جات ےگا او ی نی ےکی بی ھے میں زم کے ےن ہوا ہے رط یہ س کہ دہ زم یں آے سے لگایا 
جاۓ وہ آلہ گار یکی طرف استعا لکرنے می مطسوب ہو اک لیے اس مل مس فہا ےکر امم نے شط ا س ےک صلی صید 
کے کا رک اور جانورکوشکار پرکچھوڑ نے وا ٹ ےآ و یکا حیبہ ري اور ےکا ال ہونا ضروری کر 

وفی ظاھر الرواية الخ فرمات ہی ںکہ الد تھاٹی کے فرمان وماعلمتم من الجوارح کے فا ری م ےگ جرع 
ےن نا بت ہو تے ہیں٠‏ اس نی کہ جار جرح سےشقق ےئنس ےی ای نی کے مطابی زیکر ن ہیں اپا خر مان بار یکو 
2 کننعدہ ک ےسج و لک نیں کے جو اہی داشت اور ہے ےکا یکر نے والا ہہواوراس صصورت مم اگر چ جوارح 
کے دونوں منوں لی جرح اورکس بکا اچقا مور پا ےشن اس امتا می سکوکی منافا ت نیش ے بل لین بل ے کوک ایک 
می مراد یی ےکی صورت میں دوس ر ےس یکا احا باق تھا ء زا جب دوفوں معنو ںکومراد نے لیا گی تو لین حاصصل ہ وکیا اور ہابت 
وگ کہ شکارکی علت کے لیے اسے ڑگ یکنا شرط سے۔ 

وعن ابی یوسف تل الخ فرماتے ہی ںکہامام الو سف وای نے جوار حکوکواسب کے کن کو لک کے زیکر ن ےکی 
رط کے سے اکا کیا ےکن ایک داب دای ے جوم نے ای با نکیا س کہا ی صورت میں دوکر ےی کے مراد ہو ےکا 
۱ اغالبائ ے۔ 
گال قن اگل مِنه الکلبُ أو الَْهْد لم يَژّكُل, رن گر يك لري اَل رامق ی مايه في اة الم 


رار 9 ر اڈ ۔ شر کر 


وهو موید ہما رويتاه من حَديت عډي چ وَھُو حة على مالل کم یہ لی الشافعي ماي في لہ 


د9 


قيفي راحو ماگل گب وی وو ت اد رت ن صب يوگل ہت 


ےرم یہ مت ۳ سر 3 وو لیا عر سے 


رلانة غَلامَة الَْھَلء وَلَامَایَصیدۂ بَعَدَهُ یَصِيْرّمَعلَمَا عَلی اختلافِ الروایات ت كُما تھا في الإيِداء, 
ترجه E E ES‏ 


0 الب جلرھا EOE DNR‏ ام غار کے مان اش 
کھایا جا گاءاورفرتی دہ سے سے ہم ولال ام ٹس جیا نکر کے ہیں اور ہے ای عد یٹ سے مو بد سے ضے م خضرت ع ری یع 
عدیٹث ث سے وای کر کے ول اور ہے امام ا کک بے کے فلاف ججت ہے اور امام شالق ویش کے خلا فبھی ان ےول ریم 
ل جت سے اس د رین -ٰ 01 

اوراگر کے ےکی شکا رکیا اوران میس ےک سکھایا نچ رابک کار یس سے ال کال نے یشک کی لکھایا جات ےگا کیرک 
کھانا جج لکی علاصت سے اور بحر یں شکا رکیا ہوا جانو ر کیک سکھایا جات گا بیہا لک کہ اختلاف روایات کے مطالبقی ووم 
ہوجائۓ جیا کرو یس تم اسے یا نکر کے ہیں- 
اللَات: 

لکلب کت الفھد 4 چیا ٹا ر البازی باز شان 


شکاریی جا نوراگ رشکارٹل سے رکا لوک یاگم سے؟ 


صورت متلہ ہے س ےک راک چا سے ہے شکار یس 2 کیا نے نے شا روک سکھایا جا ےگا کا اکر باز شکار س 
کیا ےو اماپا کے گا *صاح ب کاب فرماتے ہی سک کے اور کی نز باز کےکھانے می پل اورعر مک کے ورمیان جوفرں 
ہے وددد یقت اس فرق یی ہے جوان م کے درمیان ا یلیم عم اک ا تو ہے انس لیے اس اکھانا 
اس کے خی رکم ہونے گی یل ہے اوفیعلم او کا کیا رمال س ہے ای لے ہم کے می سک ہاگ کتبا چیا شکار ل ےکا نے 
ت وکا ری ںکھایا جا گا اس کے برخلاف با زک م چوک عرف بلانے برای ک ےلوٹ ے0 
می میس اکل ےکوی فر یس ہوگا اورکھا لی کے بع کی اس کے شکا رکوکھا لیا جات ۓگگاء اور اس مت ہکی جا می رنضرت ع ری وای کی 
حدیث ےکی مون ہے جس می سآ پ ےرا ہے وان اکل ہنہ فلات اک لک اگ رکا اس ےکھا ےل م تکھا اور چوک 
اس م۲ صرف کے کےکھانے سے ھا ےکم دی گیا ہے اس لیے با ک ےکھانے سے کا رکھایا جاک ےگا۔ 

ولو انه صاد الخ سے ی ں کار یکل ب علم نے ند شکارکر کے ان ٹس ےکی سکھایا او ربچ ایک شک رکال یا و اس 
شکارٹش ےن کعایا جا ۓےگاءاوردو ارہ ج بتک ووم انت نہہوجاے اس وقتکک اک کی ہوا شیا سکھایا جا ےگا کوت 
فار میں س ےکھا سل کی دجہ سے و وکا کلپ شی رام ہوگیا سے او یلب خی ام کا شکا رکا سکھااجا تا سے 

علی اختلاف الروایات: سےاہام صاحب وو ادرتحخرات صا یر کے اقوا لکی طرف اشار کیا گیا ےی کلب کے 
لم ہونے کے ےرات این کے یہاں تن مرج ہا ںکاعد کی شرط ہے ادرا م صاحب را کے اکن ئ 


راے رم وف ے۔ 
راما الصَیوْدُ وگ اليد الي اعدم ِن قبل قا أل مها کا تر الحرم فلو هدام اة وماس بمخرز بان 
سے بر سے سب سے کات 


گان في الْمََارَةَ بان لم يَظهَرُ صَاحِبه به بعد ت بْب الحرمة فيه بالإتفاق» ومَاهو محر في بيه ۾ يحرم ند 


ر پر 


لاف هما . 


7 ا OER PES‏ رع رم ںےہ 
ترنجد: اور ہے دہ شکار جو ال نے اس سے پیل با سے ہیں تد ان میس سے ج وکیا لی کیا ال می حرمت نا رکٹ وگ یا اس 
لی ےلیٹ معدوم ے اور جو شک رفور ۶ "0 ٹس و اور ا ب کیک ال کا ما نک اس پرکاضیاب تہ ہوا ہو اس مل 
إلا تھا ق رمت ابت ہو جا ےکی اور جو ششکاراس ےک ےش ںتفوط ہوامام ائنمم وی کے ۵ 2ص 


اخلاف ے۔ 


ت٥‎ 


الد سی رک مع ےکن غار شر ہ جانور۔ جال لچلہ ہودنا قاب لکل مل ہونا -- را7 ازاہ 
طفاظت ویر وی - وا المَفاؤَپجنگل ‏ ویاد- 
پاڑے ہو شکارکی خی ن صوریں: 

مور ستل ہے س ےک کل بام ویره کے بے ہو سے ششکارکی تین ہیں او رتین میں ہیں : 

(۱) کا روچ ڑکراں کھالیا۔ 

(۴) کا رچ ڑا گیا کن وو لانیںہ بک جل می ںکہیں بڑاہواے۔ 

(۳)ششکارانمان کےگھ یٹس ہے اوراپھ کیک اے پا نیس لگا ایا ے۔ 

بین می ہیں ان یش سے ہک یکم میں حرمت ‏ فلار موی بوت تکار لوں کے شیک رکوکھا لی کی وج ے اس می کر 
مجروم ے اورگلیہی کے اخ رم تک ہکان موک وریمش بالاھاقی ومست نابول اور ترک کا ملف ز ہے 
چنا لام ر کے ھال دہ رام ے او رتحخرات صا تین سے بیہاں لال ے۔ 


پور روف 


ما قران کل س يدل على الْجَهُلٍ فیا تفده ان الْحوْقَةً تنسلیء ون فما أَحرَرَه قد أمْصّي 
الحم فيه بالإجيهاد فلاينقض : س اهاد مغْلمء ان المَقَصَودَةَ قد حَصَل بالاَرَلِء ء بخلاف غير المَحْرَزٴ 5 
وھ ن وجو لدم الإخراز فََرَمَاهاِحْباطاء وله انه ية جَهْله من 
الابَتدَاعء ن احرف لا تنسلی اَصلهاء قدا گل تین انه گان تر كه ال لاضع 1 کا للم ودل الاجِتهَاد 
قبل حص حُصول المَقْصود نه بالكل فَصَارَ دل اجهاد الْقَاضِي قبل القَصَاء. 
رجه : رات صاشان یہ فرماتے ہ ںکہ ال شکارم جو پیل ہو کا سچکعالیا جہالت پ دات کرت کیو کی کی 
حرفت بعلا وی ما ن ہےاوراس یک جس کارکو طا ری ےوک رلیاے اس می اتپا سے( عل یک )گم نافذ ہو کا سے لپا ای 
کے اجار سے وہ میں ٹو ےگا کوک تقصوداول سے حاصل ہو چکا سے برغلا ف خی رز کے کتک کی وت مقصود یل یں ہوا 
ہے اس لس ہک عدم اا زک وج سے د ہک وجصید باق ے اہنرااعقیاطا جم نے ا ےرام قر اردیدیا۔ 

ححضرت ایام م ول کی یل ہے س ےک کھان ابقداء ی سے ہل تکی علاصت ہے > کیرک فت کی اسل ف رام کی کی 


م7 اپ LE AEE DSTORE:‏ پچ 
انپ اجب ا ےکھا لی ق ردان ہوگیاکمہ ا کا نرکھا نا کم یہو ےکی وچ ہے تھا کی مکی وج ہے اوراہتم ری تبد لی حول 
قور سے پلیہ ہے ؛کیونکہ و ہکھان ےکی دجہ سے ہے ہنا ایا ہوگیا یی قضاء سے پیل تی کے اجہتبادکا برل جانا 
اللات: 
الجر پش پش اراد بمارت ادرقالیت ۔ الشیع 4ک یریی۔ 
حطرات صاب کا موقف اور ورگ : 

اٹل میں ہیا نکردو تس ری م چو تفرات ماجن بت کے بیہاں علال ہے اور ای عا تکی دمل ىہ ہ ےک گی ایی ہتا 
کانسان اپناطر یق او اپ لیم مول پا ہے اوریکھی مول چ کے خلا ف کا مکر شتا ہے اور ظا ہر کک ط رع انان ے 
بمو لکن سے اک طرح جافور وغیرہ سے بھو لکا امکان ے٢‏ ا سے جاور کے کی مرجبہشکارک پلک رکھا نے سے ہے بات لا میں . 
7 کرای نے اس سے پیل جو غا رپا ے ہیں ان سب کے تلق وہ جائل تھا اورسدھای ہوانڑی تھا : اس لیے س بکوم ام قر ار 
دے دیا جاۓء بک یہاں یناو لک کی ہوک یک ببس اس نے جوشکارکھایا ےت دہ بجو لیک رکھایا ےا شرت بجو کی وج ےکھایا 
ہےاورااس سے پیل اس نے جوشلکا کیا ھا ان میس سے مانا ال یلیم اورق می کی وج ےا اس لیے چیہ والے شکار جو شکا ری 
ےک ںتفوظط ہؤں وہ چائمز اورعلال ہؤں۔ 

22 7ئ بی ےکر خکاری نے جو شکا رتفوٹ اکر لیے میں ان سب میں ترک اک لکول مکی یا دفرار د ےکر 
عل تک گم ایا گیا ہے اب دوس ر ےکی احیارشلإ ترک لن وح کی نیا دراد د ےکر ان میس حم تک میں لگا میں کے 
کیوککہ ایک اجار اہ بل دوسرے اتاد سے یں توخا > وکل شکار ے اتراز ی قصور ہوم ے اور یتسود پیل اجار ے 
اک ہو چا نت 

اس کے برخلاف نی محرز اور رکفو شکار میں چوک رقص وو ہی ماس لیس ہونا ہے اس لیے جل یس بپڑے ہو اود غی رہم 
دست شکارکو ھم ےتا مقر ارد یدیا تاک جانپ م تکوت پیا مال ہو جاۓ۔ ) 

ولەالخ خضرت امام اعم مشو کی وکل ہے ےک جب ایک مرجب افو رکو اسای ورس رصا د گیا تز اب پیش میٹ کے لیے 
کا رک کے اسے نکھانا ا کی فطرت اور جبلت ب کی او راکرد ہکھا لیا ےا ہے با کک م لآ نی ےکا کک مکٹروراور نان کی ء 
اپ ای کےکھا ےکوش روخ بی سے بات اور حدم تیم و ل کر ی گے اور جب ووک ںکھا ےگ او ایل گ ےکا کا یگ ھا 
ہے اس لیے و وکیا کھار ہا ہےء اور اس کے پگڑے ہو ئۓ تما شکارترام اور نا چان ہوں گے خوادد رز ہوں یا خی رز کیونکحرفت اور 
تی مکی اسل بھی بھی فرامؤ نی کی جائی ال لے اس کےکھانےکونسیان اور شدرتِ جوم کس بک جہالت اورعد نیم ول 
می کے 

وتبدل الاجتھاد الخ جخرات صا جن پیا نے اچاد ونر کی جو بات ہے یہاں سے ا کی ترد رک ے ہو سے 
صاحب پرا یر مات ہی ںک صو رت م لہ می لآ پ کا اجنتبادکی غلط ہے کوت ہآ پ نے ارا تور بنا ک اہتنا دکیا ے ج بک شکا رک 
مق اراز و ےاوراکل سے یل پیل اکر اجتا وس تیر بی ہوجائے فو ردرست اور ہا اوا ی سے پیل اجتا رکا حم 


EE‏ ر ہجو ر مر 
ساقط ہوجا کے گا انز اصورتت ستل یں نسیان اور شرت جو وسا ئے رک کر عل کا چو اہنت کیا گیا ے٠‏ عد لم اور ہل تکی و 
سے وہ مہا وسا قط ہو چا ےگا اور شکار رز یں کی رمت ب یکا شھوت ہوگاء ا سکیا مقا ل یں ےک کی سک می تقاضی نے اجتچا دکیا 
اوراجتہا و ے وو کی تع ب نی کان پرا ے فیس کو ری اور یکل دی سے بے کی اا کا اہجتچاد بد گیا اور ای کے جن میں 
کوئی دوس را فیصلہاورع مآ گیا تو اکا پہلا اجنتماد اور ای اناد سے ثابت ہے دالا ساط وجا ے8 اور وو ا اچتا وت لِ تول 
ہوگاء ای طرح عصورت ستل ںی ہلا جیا را قط ہو جا ےگا اور ووسر اتی مول ہوا 


ہہ ۶چ ا گ ہے GI‏ ل کا“ .- مود سی 7ڑ بجهله 
ولو أن صقرا قر مِنْ صَاجبه قَمَكتَ جين تم صَاد دیو گل صد نه ترك ما PRETTY‏ 
کالگلب إا گل مِن الصيد. 


رنجد: اورا رمک رو اپنے ا کک کے پاس سے بھا کا رعو ی دمم رکر اس نے شکارکیا و ا کا شک نمی کھایا جا ےک کیو 
ای نے دای پچ زچھوڑ وی سکی وج ےم یفن ہوتا ہے اپا ای کے چائل ہو ےکا فیصلہکردیا جا ےگا جی ےکا جب شکار یں 
سےکھا لے۔ 

صقر )کہ افر )رار مکی بدا کگیا۔ امک )رار ۔ 
بوڈ سے شکارىی جانو رکاج م: 

مورت ستل ہے ےک ہاگ کوٹ شکرہ اپنے مالک کے پال سے اکر بھا گیا اود ال کے بلانے بر دہ لو کن ںآیا کر 
ھا گے ےکی وہ بحا نےکوئی شیا رک ا عم یہ ج ےکا کا رٹکیا جا ےگا *کیوکہ ما نک کے ارا کر نے جا ای کے 
بونے پر واک ںآ کے سے ی کر لم اونلیم یا قراردیا ا تاہنگر چکگ ال نے ایا کی کیا اود بلانے پر دہ دای نی ںآ یااس لے 
دہ نم یاف تراد پا ےگا اورا یکا شکارترام ہوگا جیے اگ رکما شکار مل سے پک نے تو کی خیرم مقر دی جا ےگا اور کا 


شکار کی تام ہوگا۔ 

رید ےا ےر و و یی ”52 امک ید و ےر ےھ ور 3 دھ 
وو شرب للب من ڌم الصَیْدِ وَلَم اکل من اكل لاہ مُمْيكٔ لِلصیِْ عَلیهء وَهھٰذا مِنْ عَایة علمه عَیْثُ 
شرب فَالَايَصُلمٌ لصاجبہ وَأَمْمَكَ عَليه مَايَصُلَخ 1ا . 


مم : او را ر کے نے کا رکا خون بی یا کان یار سے پش سکھا کا رکوکھاا جا ےگا ال نیےکہدہ ماک کے لیے 
کا رورو کے والا سے اور ہے کے کی قاس مم کہا نے امک زی ہے جوا کے مالک ےکا م کے انیس ہے اور جد چ ای 
جن کے ات ی ل 

اللات: 

۱ کلب اء درندہ۔ دم چون , - مسك رو والا شرب پگیا۔ 


و انال جلرزم) AREA PIER‏ اکا م شگار ہے بان ٹن ۲ 


تاا رر فخون پی نے کم ے؟ 
ستل یہ ےک اگ رس یکاپ مصلم نے کا رک کے اس کے خو نکو پیا اورگوشت وخ وکو پا تج یس لگایا م ہے س کہا کا یہ 


شکارعطالل اورطیب سے کوت کے نے جو پیا ہے شی خون ودم تک کے یکا مک یں ہے اور ج ما نک کےکا مکی چ ےیکت 
هه 
ارد ےرکاے۔ 

ول اع الصَیْد یِنَالمَلُم ثم َع مه قطعة رأف ای ری کل يوگل مابقيء لته لم ق صي سيدا قَصَارَ گم 


تو 


1 ت 2 f‏ سے ایی 1 
اذا ای رت طعا یرک ردا 5ا و الک اح ر ر ر مِنهء لان ماگل مِنَ الصَيدء رَالشر 


ہو 


س,. ےر ح ےت ل و ہو ود ب 2 3 س 


ترك اکل من الصَيْدِ فَضَارَ گما ِا رَس شَاتَکہ پعلافِ مَاڈا قعل ذلك قَبْل أن يَُْرِرَۂ امَك نه 


تنجد: اوراگرشکاری کحم سے شکارک نے لیا نچھراس میں سے ای ےک ڑا کا کرک کی طرف ڈ الد یا اور کے نے اے 
کا لیا تو ماش یکوکھایا جات ےگا کیرک وہ شکا رکیل ر گیا لپا ہے ایا گیا کے کا ری نے شکار کے علادہ دوس اکھانا سک کی طرف ڈ الا وہ 
اورا ہے ہی جب کے نے جملا یک کر ما کک سے شکار تےکر ا ےکھالیا ہکوہ اس نے کار یل ےکی ںکھایا سے اور شکار بیس سے 
کھان ےکوجچھوڑ نا بی حشرط ہے ءابذرابی ایا وکیا یس کے نے شکار ی کی بر یکو پھاڑکھایا ہوہ برخلاف اس ورت کے جب مالک کے 
ا از سے پیل کے نے یت کم کیا ہو »کوک ای می شکار ہو ےکی جبت با ہے۔ 
اللغأث: 
لإقطعة کا وئب 4 لاک ا ۔ طافترس 2 کیا وشا کرک ۔ بحر زہ) ا ا وکفو اک نے۔ 

شکار ل اکرو ی کے بح دکھا ےو اک عم : 

مورت مستلہ یہ س کاک کی کا ری نے شک رکردہ انو رکوکلپ مملم سے ےے لی اور بچھراس چا تور میں ےکوی کا کا کر 
سک کی طرف یکا سے کے ےکھا لیا تو ال سے بای ھا رک حلت اوراباحت کو آ ںآ ےکی ءکبوکنہ جب کے نے شک رکو 
کر با کک کے جوا لن کروی تو ا کا اعم وکیا اور ما نک کے نے لی کیا وجہ سے وہ شکار شکار کے زمرے سے نار گیا ءلپفرا 
شش ر کے کے لے اس کار کے علادہ دوسری چزرکھانا ملل ہے اہیے بی اس کار میں ےمان کی علال اور چا کر ہےء ای لیے 
و کرای یاس کر اکر با کک کے جال ےکر نے کے بعد با کک کے د سے لی را زخو کا پچھلا نگ کرای شکارٹس سے ہکا لے 
بھی بھی ہیں عابت اوراباحت برق ارد ےکی ہرگ اپا حتت کے لیے کت کاشکا رٹ سے نکھا ناش رط تھا اور وہ یہاں موجود ے حن 
کے نے شکارٹس ےی سکھایا ےہ بلک ما نک کے ہت میس جو چ رز ادرتفوط ہو یھی ا ےکھایا ہے اپا ی رع ما کک کے 
اج کی در چیکھا نے سے ال نکی حعلت اور ابا حت می کو کی فر کی ںآ ا ای ط رع برکورہ شکار ک ےکھھانے ےکی ای کی حل اور 


لم ناسل بلر) RETAINED‏ اکا م شکار کے بیان کن € 
ا حت می لکوئی خر کدں وکا اور کے اگ ہکن ما کک کی کر یکو پاک رکھا ے نے ےا کی ہا کی علا میں ہوگی ای طرع مالک 
کے ات میں موجود شک رکو چان کک رکھان کی اس کے لکی ملام یں موی اور شی علا رہ ےگا۔ 

بخلاف الخ ال کا ماگل یہ ےک ہاگ شا کوشا رک کے جوا سن ےکر نے اور کا رک کے اےتفوظ وگ کر نے سے پیل ہی 
کا ای کار یں ےکھا نے نو اب بای کا کھانا علال اور ہا زی ہہوگا یرتک ام از اورحفظ سے پیل اس خکا ر ا 
ہت باق ہے لہفرااس حال می لکھانا شکا رک ےکی عاات ‏ سکھان ےکی ط رع ہے اور کا کر ےکی حاات میں اگ رکا شکار یل سے 
ھا کے تو دعلا یں ہوتا ءالرااس عالت شی کھانے ےکی شک رعلا کی ہوگا۔ 


6 دے 2ے ہے کو کے ا۔م اہ sf‏ ور ا ر 


ولو نهس الصيد فطع مده بضَعَة قاگلھا ثم اذرك الصید فَقَتلهُ ولم اكل منه لم يوگل 


جاه حَيْتُ اگل مِنَ لصي 
وید : ورگ شکار پیا اورا سے ای یک ڑا کا لکر اس ےکھالیابچھ رشکا رک وپ کر ا سے مارڈ الا اور ای میں ےکا تو 
( بھی ) شکا ری مایا جا ےگا ءکیونکہ ہے چائل کے کا کار ہے؛ ال لے کم کت نے شکا ریش سےکھالیا سے۔ 
اللفاٹ: ' 
ازس 4 جنا لإبضعة حص مگڑا۔ ادر ك ہہ جالیا۔ 


شکارترام ہو ےک ایک صصورت : 
مورت متلہ ہے س ےک اکر کی ی نے مھا اک کی کک وار کے لیے روان کی او رکا کا رکو رک ھک اس ب جحیٹ پا 


لین بو راا رای کے تیآ یا لہ شکارکا ای یک ڑا کی کر کے کے بات لگا ےا سکیا لی چلرکھانے سے فا رف موک راس نے 
اس ششکارکو یلرک راے ماردیا اور ای م رحب رای میں ےکی سکھایا ت ا کا عم ہے س کہ وہ کا ر حرام اور نا انز سے او را کا کھانا علال 
نیس ہے کیوککہ جب اولي وہلہ ہی یش اس نے شکارکوکھا لیا و کھانا ال کے اب ہو ےکی دعل ب نگئیء نذا بعد میس اس کے 
توف ہے اور ہکھانے سے الک ایا ہوا شکار علا لال ہوگا_ 


g2‏ 0 7 دی ےڈ 


صید کلب 


ار سی و وس E E‏ 


go‏ ےگ و 


الصيدءرلانة لو او گل هِنْ تفس الصَيْدِ في هه الْحَالّة لم یضر دا ك ل ما او وا شا 


کے کے ۔ 


اوی بخلاف لوج الأوّلء لذن اگل في حال الاصطیادِ فَگانَ جاھلا مم گا لتفیه» وَلا‌نَ نَهُس البضعَة 
قد ر لال وذ بكرن جيه في الاصْطادِ ديشت يقي اة من يدرگ اول قبل اذ يذل 
لی الوجہ اول َبمْدۂ على الہ الثاني فَل يدل على جَهُله. 

تک : اورا کے نے جیٹ ہو ۓےگکڑ ےک بین ککرشکا رکا بھی کیا اور اسے مارڈالا اور ای نیل س ےکعای کی اورشکا رکو ای کے 


کس 


1 ایا بل SIOR‏ ری یا اب اام ر کے مان ا 
الک نے نے لیا پچ رکنا ا کے کے پاس س ےگ اور ا ےکھا لیات شکارکھایا جا ۓگگا کین اکر اس حالت م راغسں یر ےکھا 
تا کی نقصان دونہہوت لو جب اس نے ار سے جداکڑاکھایاادردہلککڑاہ اس کے ما نک کے یےعلا ل یکل ہاو بدرجۂ اول 
شکارعطال ہوگا_ 

برغلا ف بی صورت کے SEE RSS EEE E‏ 
رو کے دالا ہوگاءاوراس ل کک ےکا بھپنا بھی اس لیے ہوتا ےا اک ہکا ےکھا نے او ری نے کار میں حیلہ کے لیے ہوتا سے یڑا 
کٹ ےکی سر شاکرپ نے ادن کا نے کے سن کان وت نل موک ریھڈ نے کے بع کھا 
دوس ری تصورت ب وکل موگاء ای E‏ چات پروی لکئیں ہوگا_۔ 
اللغات: 

27 س ب گوشت کا لکر یا نور ےک رکھانا 0" »حص درك پلا 2 پچنا۔ بان چ جرا ہواء کہ ہ ہوا۔ 
فَاحیلةچطریتہ پال۔ 
کماشکارلا نے کے بعد با میا ہواکھا نے فو اکم : 

مورت متلہ ےس ےک کے نے شکار کے سکوی عض وکا نا لیکن ا ےکھایا ہیں بک اس پوت ککر شکار کے جک ےن کیا اور 
ا ےک کہ مارڈالا اورپ سابقی یہا ںچھی اس نے شکار مس ےک ںکھایاء بک الم ا ا ت 
لیے ذرکورہ شک رکوکھانا علال اور چا کک ے اگر چہ بعدمیش چ اکر ہیی ہو ۓےگکڑ ےک وکا اٹاک رکھاانےء ای لے ےک شک رک با کک کے 
وا ےکر نے کے بد جب خو شکار بش سےکھانا کت کے لیے چا کڈ اورمباح سے نے چم ہم ہوم ےکر ےک ھا نا بد“ ادلی علال 
ہوگا کوک ڑا ما کک کے علا ل یں ےب پرا کے کے لیے ا سک اکھا نا بد رج“ وی علال ہھگا۔ 

اس کے برقلا ف کی صورت بیں جو ہم نے شک رکی تم یکا فص ہکیا ہے وہ اس وجہ سے س کہ دال کے نے ھا رک ےکی 
مارت ٹیل ہی اس ےکھالیا ے اس لیے ال مرکم تک بفیاد ہے کے کو جائل اوراپنے لیے کا رک نے اوررو کے والا رار وی کے او رظاہر 
ےک جب کے م تل مکی صت حدم ہو جا ےگ را ںکاشگارعلا لس موی ' 

ولأن الخ ا کا عا کل بی ےک کے ویر ہکا شکار ےکی ع ےکوٹو چنا اور تپا دوط رح ہوتا ہے(ا )کھانے کے لیے )٣(‏ 

کا رک رکز رک رن ےک کے ساف اسے چا نے کے لے ؛ ا ب اگ ری صورت ونکت کا رونو کر کا ڑاکرانے گنز بات 

کی علامت ہوگ یک کے نے اپنے لے شک رکیا سے اب اوہ شکارترام موک او راکرد ورک سورت موق فو پپنے کے اع کار کے کے کا 
ا ے اوراے یکر ما لک اود ھکار کے خا کرد ےا یا با تک دیل ہوک رک کے نے ما کک کے یی شک کیا ہے لپذرا اس 
6 رککھاا علال اورمباجع ہوگاء اورک نے اور ا تک کے ہو ان ےکرنے کے بعد کے کا کھانا ا سکی جالت ولش ہوگا۔ 


د س در یا سے رمد ٤و‏ وی ہد j‏ 


لان ون اد انر یل الکن تحت غا ان لا وان ن تد کا سی مات کے بر گل ء وَکذا 


FE سوہ ور ود کر رد ود‎ CE oC 


لازي وَالسَهُمٌ لن قد على صل قبل حُصُوْلِ لقصو بالیڈلِ, اذ المَفَصوَد وَهَو الابَاحَة ولم بْب ٰ 


و اپاپ جلر(م) EOE PIER‏ اک م غار کے جیا ن س م 
0 ا ہو تج ھشرجت 


کول زززل شیپ ملق فا یز لی اش قر کته ا ران دہز ل 


سے سے 


الاستعمَالء وجه الطًا انه قد اعارا ل کت يد ا الْمَذبَ ائھ مَقَام ال الب . 
ر فو الہ فار مر بح وهو ائم ام التمحنِ من البح إذ لا 


5 ع (E‏ سو یں دج سے و۶ 
من عبار لانه لابدله من مء رالناس ارتو رن نها علی عشب تاره الس والبتاَۃ ف 


مر الح ادير الحم على مَادَكْرنَاة. ۱ 

اشنم : فماتے ہی ںک ہاگ ارسا لکرنے وانے نے شکارکوزندہ پالیا و اس پر ای شک رکز )کنا واجب ہے او راگ راس نے ف 
کور کفکردیا یہا لک کک شکارم گیا اس ےکھایا ننس جات گا اور ا بے بی باز او تیر ہے ؛کیوکلہ وہ بدل کے ذر بی قصو رکو س سل 
کھرنے سے پیل اکل قاد موی ہےاس لی ہک ابا حت :یصو و ہے اورشکارکی موت سے پیل ابات شاب ت نیس موی لپ اہر کا 
م پل ہوجا ےگا اوز کم ال وقت سے جب مرل ال شکار کے ن قاور مو کن اکر گار ای کے پاتھ یل مو اور وہ ای کے 

ذنا را در ہواورای شش بویع اور سے زیادوزندگی با و ظا ہر وہ ا سے کا ا ےگا 

۱ عطرات ین ےڑا سے مرو س ےکر دوعلال ہے او بجی امام شاف وی کا قول ے :یوک مرسل اسل پ قاری ہوا تہ 
ایا وا اہی ےتلم نے انید یھ اور وہ ای کے استحال قا درکیں ہواء ظا رال روا یکی ول ہے ےک وو انارک طور پرقادر 
وکیا کی وکل ف نبرا کا ہمت ہو کا ہے اور تہ رت لی ال کے ام مقام ہےء اس ل ےکا کا اتبا نہیں ے, 
ونای کے لیے ایک برت درکار ےء اور ڈ نی کے محال میں ۲ہارت دہدایت کے متفاوت ہو ےکی وجہ سے اس مت بھی 
رفاوت ہیں ء انح کا حدارای تہ ہوگا ےم نے جیا نکیاے۔ ۱ : 
اللغاث: 
۱ حي( زندہ۔ ند کب ةذ نرا اکر ۔ اسم تیر الکن ترت اطا عت کت 0ك سَ4 
۱ ری بارت اد ا ادارا کی ہے 
زت دہ شکار ل چا کےا ےڈ کنا ضروری ے: 

و رر تل یے ےک اکر ٠‏ نے کت یاباز دی روکوسکھا اورس رس اکر شکار کے لے کیا اوراس نے شک رکیا اب اکر کار 
مرجاجا ےو ا سکاکھانا علا ل ہے او رارضا ردو کر ما کک اورم رہل کے پات جانا ےت پچ رذ کے !خی را ےکھانا علا کیل 
ہے اورعلت کے لیے ا کوؤ ن کر نا ضمردرکی ہے »رٹک بیہاں اصل اور دل دولوں چ زی جع ہیں ین چانو ر ےوش کی عل میں 
اکل ےس کاس ےش ری ریت پر ذ کر کے ی اخقتیارکی کے بحدکھایا جاۓ اور برل ہے سی ہک کے ادر با زک کچ وقت یہہ بڑ کر 
زا گی سے چانورکوطا لکیاجاے اور اہر ےک جہاں اسل بترت ہوئی سے وہاں بد کا عم ساط وجاجا ے اور ورت 


ر فا Ee SAFER DIL‏ 
مل مل جک شکاری اور مل نے زندہ چا ور پک ایل مت زم اخزیارکی پرفدرت اک لکرل ہے٤‏ اس ےی ےک ششک رکا مقر " 
اباحت ہے اور انو رک موت سے پیل ابا حت ای کٹ موی اور چوکہ چا نور زدہ ےء اس لیے اب جانورکی علت کے لیے ا سے 
ذ کرنا ضروربی س لبو ضابط ج ”الأصل أن من حصل على الأصل قبل حصول المقصود بالبدل یرجع الحکم 
لی الأصل'“ ین جوش برل کے ذ رب قصووی س لکرنے سے پیل بدل قاد ہ٠‏ جائۓ اس کون می عم اص لکی طر فعورکر 
ےگا ءاسی حطر صور رت متا می ںاھ یحم ال مین و اخقیار کی طرف کو دک رآ ےگا اور رون ذ نع جانو رعلا ل ئل ہوگا_ 

وهذ الخ فرماتے می ںکراوپہ جم نے بدو ف شکارکی مرم عل کم میا نکیا ہے دہ ال صصورت میں سے جب شکارکی 
کار ےن قاد ہواوراسں کے پا چ ری دی رہم دست ادرو سکوئی رکاوٹ نہ ہو یں ای وچ ے مکل اورشکاری 
کوؤع بد دت نہ ہو2 ا ورت میں حرا ین ہلت کے یہاں د کا م ساقط ہو جا ےک اور یدو ذ ن چاو رال ہوگا 
ام شاق می بھی ای کے وای ہیں »کیت جب ون و قاد ہوا وگو ی وو کل می پرقادرکیش ہوک اور ظا ہر کہ جب 
ال برقدرت تہ ہوئی تو تقصودکو پرل اور ناب کے ر ع عاص٥‏ کیا جات ۓگ اور ڈت اطاری بی سے بی شکا رک حلت مامت 
ہوجاۓ :یی ےکم اکر پا یکو دکچھ نے ال کے استعال پرقادرنہ موتو اس ےکن می بھی بی یم اتل من وض کی طر فہوزہیں 
کرتاء ہکوہ اچ جم پہ تراد تا ہے اک طرع یہا ںبھ یحم اکل سی ذ مع اخقیار کی طرف کو سک ےگا بک ناب ےکم 
بل جا ۓگا۔ : 

ال کے برخلاف اہ رالروا یکا فیصلہ یہ ےک اکر چا لور ٹل اتی حیات ہدوہ کردہ جانور سے زیادہز نگ سو کر ہو 
و پھر برون ف اک اکھانا علا لکیل واد مکی فن پر قاد ہو یا نہ ہو ال لی ےک زع نیقی تر رت کے تلق لوو ںکااختلاف 
ے اور رذن کے تلق ارت اورم کی ےکی مات ف ن کے جوا لے 3 میں ناوت ذا نے شکار کے 
کار کے اھ یٹس جا ےکوفر رت ٦ی‏ ال نأ کے ام متام انا ہے او رورت مستل ہل وگ مکی او رخا ری کے قضہ شس شا رآ چک 
ےا یے وو سکم ذ زگ قاد رارک جا لگا اور بدو ڈ نای کے لے کور ہ شک رلوکھانا علا ل یں ہوگا_۔ 


ا 


٭ خر گج سس ٭ ‏ ھ و ارام کی وہر ر £ زت 2 اص سس کا ےو روص و 
پیِتلافِ مَا إا قي فيو مِنَ اليا معل ما قى في الدبو ح»رلانه ميت حكماء الا ترى أنه لو وَقع في الّمَاءِ 


رر رو ےر ک8 کو رد وڈ ےر ا ر س 9 روید و و ہے سو وھ 7 i‏ وگ روہ 
وهو بھڑہ الحالة لم يحرم كما إذا وقع وهو ميت» وَالمیت ليس یِمَذیٔج وَفصل بعضهم فيو تفصیلا وهو 
4 بر ور شا ہج سح کے ہو وڑوے 5 9 ر ے2 ہو وو ڈ5 ے2 ہہ ۴ ا 
اه َم يمن لفق اة لم گل وان لم يمن لضي لوف لم يوگل عنةتا خاد لاف بای ء 
ٹاو ے ہے 2ے صو ہوے۔ ت ا ہس ہے اط 7- سے َ‫ 
لن لاَق في يده تم يق صدا ڪل حم دا اللاضْطِرَارِء وها ا گان بوهم باه أا دا َو بط 
سر سو رہ رید ہب O‏ ت و یں 2 بے و ٹر ود سس درو ہے dr sgt‏ 
واخرج مافی ثم وقع في ي ضاجبه حل لان ما بقي اإضطراب المذبوح فلا يعبر كما إذا وفعت شاة في 
پر دہ اہی رہ f‏ کے ت ص >> کے 7ھ ی ہے۔ ت 
لمَاٍ بعد ما َء وقيل هڏا فولهُماء اما عند آبي حَييفة موي يوگل ضا رنه وَقَع في دہ حي 


ا ت 


ا 7 وو 2 اہ ڈو پے ص ت ا 2 و او نے ۱ 
فاد الا بذ كاة الاأختیا: ٠‏ ڈا الہ المع دة ان الله 
بحل إلا بذ كاة الامحتیًار ردا إلى المعر ية على مَا نذ كرة إن سَاءَ الله تعَالى . 


= 


سے 


2 ہے رھ LOSER OST‏ اکا م تار کے پان جج 
نی : لاف اس سورت کے جب عار ریش اتی زندگی باقی موی نم ہو مس ہا رک سے اس ل ےک و وکا مراہوا سے کیا 
و کے بی کار شکار إل سے اوروم ای عالت پر ہو را میں ہگ کے اکر شکار 7 سرا اور وو مرگ اول 2 
یں ے اور حف رات نے ال س نمی لی ے ادر دہ ہے ےکر اکر شکار یآ فق د ہو کی وجرے ز٤‏ ا رر مولو اے' 
نمو سکھایا جا ےگا اوراگ یع وق تکی و سے نا قاد تہ ہو مار ے یہا ں لکھایا جا ےگا ام شای وی کا اتتلاف سے 
کتک جب وہ خا ری کے ات می ںآ گیا تو کا رکیں ر گیا اپا کات اضطراریی امم پال ہ وکیا اود ہے اک ورت یل سے جب شکار 
کی بتاک م ہو کین ار کے نے اس کے پیی ٹکو ییا کر اس میں جو ھی تیا ا سے نکال لیا روہ با کک کے مہ سگیا تو عطالی ہے٠‏ 
کیوہاب جو با ہے د وھ بو جع کا اشطراب ہے اپ زا ا کا اختپارکٹس ہوگا کے ذ ن کے جانے کے بحدرکو ی ری پا یلگ رجا - 
او دکہا گی کہ خضرت صا تی کا ٹول ے اور امام ابوطیذہ لٹ کے ہاں ہیک یکو ںکھایا جات ےگا ال لے کو مکار ما کک 

کے پات میس زندہ پچ کیا ہےء اپا ن اقتا ری کے بخ روہ علا لیس ہوگاءمتردبہ تیا ںکرتے ہو سے جلی ا ک کم انشاء انش تال 
اسے یا کہ سس گے- 

منہج( ن گل لذ کا ہا کے۔ اضبق گی ۔ [فقد ہکم ہونا د ہونا۔ لالم یعمکن )تدر ت نیس 
ہوئی۔ پھر ڈیة چ بلندکی ےک کرم نے والا چانور_ 
اکر جا ور یش صرف م ہوںح چانو ری زق بان ہوٹے ا یکم 

مورت متلہ یہ س ےک اکر شیا کردہ انور سم زندگ یک ر بورح انور سے زیادہ ہو بای کے برای ہوقذ اس صورت 
ٹیس ا بھی شرا بے بوح قر ار وی کے اور کا تی اط رارک بی سے ا لک علت ثابت ہوجات ےکی اور بعد یں اسے فع ںکرنا 
پڑ ےگا ءا ل ےک ہے جا و رما مر چا ے اور را سیل اک شیل بقااۓ حیام تکا نوہ زٹمکا ورو ےیک وج ے شا رط ری اور 
بے ین ہے اورجشس طرح ذ کے بعد نم بد تا ہے ای رع دہ ت پ د | ہے اور چوکہ ن بوح علا ہے لہا یک علال موا 
بجی وج ےک اکر وہ کا رای عالت شل پان یں گر پا ےو بھی دو علال بی ر ےگا میں ہوگا جیے اگ رمراہواشکار ہا نے بوخ شکار 
ا جاور پان یش چلا جا تو ووی صلا ل ی د ہتا ےرام یں ہوتاء اک طرع پرکورہ شا ری علال ہوک اور ا سے ماما مرر وق رار ریا 
جا ےگا اورمردہ چولکہ ذ ع کا لیس ر چنا ال لے اس می ںبھی دوبارہذ کی ماج ت نیل موی _ 

وفصل بعضهم الخ ا کا اکل ےس کاک کے وی رہ کے ششکا رکز یکر نے کے بح دای میں ای زندگی ہو جوڈ جح اکرو 
جا ری حیات سے زیادہ ہو ال صورت میس حرا ست مشار شکارکی علت او رمرم ملت کے تخل فی لکرتے ہیں ء چنا نر اے 
ہی سک گر شکار آل ون سی تچ رىی ویر کے نہ ہو ےکی وج سے ذ نع قاد تہ موتو اس صورت ٹیل شکارعطا لی ہوک یوت اس 
صورت بی عدم ق رت پر جوکوتا کی ہے دہ خو وشا ری اورارسما کر نے دا ےکی طرف سے ہے اس لیے یہاں ذکا ة اششطراربی سے 
طت اب ہو اوراگ رن يعدم قت وق یی کی کے او راز یکن کر امت ی دل غا پوو ا ضورت 


7 اب بلر) EATEN FIER‏ اام شکار کے مان شس ٤‏ 
می بھی مار ے بیہاں دہ غار سکھایا جا ۓگا چ بکامام شا فی بلط وغیرہ کے یہا ںکھایا جات ےگا کیرک جب زی برعدم لد رلک 
) کی عل ی ونت ےن اہر ےکہ ذ نع احقیاری ق درت مسل یں موی اس لیے ذکاتہ اشطراری ہی اس انورک عل تکا سیب 
وی اورای سے ا سے صلا ل رار دیا جا ےگا۔ 

وهذا الخ فرماے ہی ںکہ مائل میں با نکر دہ ھار یبمل ال وت ہے جب یہ بات م رک ممکودہ ٹم سے چان رمر ےگا 
یں اور وہ زندہ بچار ےگا مان اکر رن الب م وکال زنم سے ذہ جافورم رجات ےگا او ال صورت یس سب کے یہاں زکات 
۱ فرارکی ی ا کی علت کے ےکا ہوگی اوراسے دوباروڈ نی کر پڑےگا۔ 

ھا ذا الخ ا کا عامصل یہ ےک اگ کار کے کا زم اتا خط ناک اور زور دار ہوک شا رکی حا تک کو تح وش 
کت نے اس شکا رکا نیٹ پھاکرا کی آ شت ویر با رکال دی چواوراکی عالت م ووا کک کول جا ے و اس ورت ٹیل وہ شکار 
علال ہوگا اور ا کی علت کے لیے زا دی اور ذکا تی انار یکی حاجم یں موک »وتک پیٹ دقیرہ پھاڑنے کے بح داب ای 
کار یش جوحیات سے دہ نک مکا ا تما اورور کا اقطراب ہے اور ظا ہر ےکہمرنے سے ملاو شکاراور چاو ر وتر وکو ڑا بہت تا بے 
ضرور ہیں اس ے اس تڈپ اور اطرا بکا اتپا رکں ہوک جی اگ رذن کے جانے کے بح کو یک ری پا نی می کرجا اور نے گے 
ای نڑ پکی وچس ا بر یکو زد ارد ےکر دوباروال کے ونع کا می ا جا ےگا ءاسی طرح صورت منلہ می بھی کت ۱ 
ازم ذکا تی ا طرا ری ب نکر شک رکی الست کے ےکا ہے ءلبرادوبادہ اسے ذ کہ ےکی چچندال ضرور ت کیل ہے۔ 

وقیل الخ امام ابویک جصاص را زک فرماتے ہی ںکہاوبہ ییا کرو ایل رات صا دن کا تول اور کک ہے ور تل امام 
ام ول کے ہاں اس ورت می کی کات اقتا ری کے بخیر وہ شکار علا ل ہیں ہوگا > کوک جب دہ غار مال کو زنر وی گی و 

کاٹس ر وکیا ال سل کہا یکی علت کے لیے ذکامتت افیا ری ضروری سے جیے رکوک چان و رکتومیں میلک جائۓ بای بلب زین 

ےکر جاۓ اور زندوئل جائے تو ا سکا مکنا یا گرا 2 ت اختیاری ضروری ے» اک طرجح صورت 
مکی تر ہم رست ہونے وا نے کا ریاعلت کے لے وکات اخقتیاری ضروری ہوگی اور ای کے غیرد علا ینیل ہوگا_ 


هدا لذي دَكرناہ اذا ترك ال یه فلو ان داه حل اكه عند أي حَییْقة داي ء وَگذا الَمترَذَِة 
بت یشسسش طت وولو و رٹ و تى لا 


و ہو ے > 3 ود 


ذكيتم4 (سورة المائدة :۳ اِستَاهُ مُطلقَامِنْ عَير فَصُلء وعند اي يوست مايه ِا کان بکالٍ امیش 
درا : سے عو 7٦‏ 7 2 7 
و لاو ته لم گن مته بالذیٔحء وگال مُحَمَد مح بای ون گا وی ملا رق تا تل اذز 2 


کے نکاس کہ و دسر 


7 وا قلا نه ل٦مُعتَرَ‏ بهذو الَْیاة على مَاقَرَنَاه. 
زچه: جو و سج شی و کت 
امام ابوحزیفہ وشو کے یہاں ا ارگ لال ہے اور ہی ی د افو چھا پر ےگ رکرمرجائے اوردہ چا جوددسرے جاورکی یاک 


5 نال جلر(۴) LOGAN SPIER‏ اجام تکار کے بین مل 2 
سے مرجاۓ اور وہ جاور جا کی مار سے مرا ہو اور وہ چاو ری کے پپی فک و کے نے بپھاڑ وی ہو اوراس میں حیات خطیقہ با 
حیا ست ظاہرہ مو چوو ہو اوراک فة کی سے ای سل کہ الد تال نے ”الا ما ذ کیہ“ فرما کرب کو لفصیل ےق شش کیا نع 

اورامام ابو لوسف وشیا کے م000 اک رشکارایکی عالت پہ ھک ہا ل جیما Ea‏ نے 
کیک ا کی موت ون ےکی موی ہے امام مد یھو رما تے ہی کاک اس جعیما شکار ون کر رہ الور سے زیادہ نو رہ سکتاہونو 
علال ہے ور نکاس »یوک اس زوک یکول اتپا رکیں سے جیا بت کیاے۔ 
اللغاث: ۱ 
الت ڑ کی ون کن المتریة بانری ےگ ے والا rT‏ 
گے سے بلاک ہو۔ پالم فة وہ جانور جو رای کے سے مرا ہو کچ اڑا الذئب 4 بھیٹریا۔ 
ڈنک نے سے پر طورعلال ہو جات گا: 

صاحب پدا یف ماتے ہی کہم نے ادپر جو امام ابوگررازکی کے دوا سے سےا ام صاحب اورتقرات صا ٹن کا اخلاف میان 
از ون رت کن سے جب زی نے ان جا کو کا ون رای تے نے کرو رحب اور 
صا ٹین تا سب کے بیہای ا کا کھانا علال اور چا ہوگا_ 

وکذا المتردیة الخ فرباتے ہی ںکہ جم فا رک سے دب یع مترد یہ الہ اورموقوذ وی ہکا بھی ےک اما مام ویو کے 
یہاں بدو ذ پان میں عل تآ ںآ ےکی خواہ ان ٹیس حا ت نہ ہو یا یات ا وره جات خفیہ سے مراد ہے ےک اس سے جاور 
کے زندہ ہو کاعلم ہوجاۓ اور جات تلا چرہ ہے ہےکہذ کرد جا ورکی حیات سے زیادہ حیات ہوہ بہرعال امام ام وو کے 
یہاں لت کے لیے ان س سے ہرم میس ضروری ہے یوگ ال تعاٹی نے می الا طلاق ”إلا ماذ کیعم“ فر مایا سے اورال شس 
جیا خخیہ اور حیات نا مرو یکو لصب ل یں کی ےءاس لیے امہ ان میں ےکوئی جا فور زندہ ماما ے نے ا ںکی صلی کے لیے ذ رکا 
اختا ری ضرو ری ے گویا امام صاحب لٹ کے یہاں ممترد ویر ہک عل تکا ارڈ اور ذکات پر ےی زندویل ہا ےک ورت 
مذ رد ری ہے خواہ حیات تا مرہ ہو یا حیات خحلیہہ جن بک ترات صا یی کے یہاں حیات برحل تکا رار ہے چنا امام 
اولوف وی کے ہاں اکر وہ چا نورا بز میس م رک اس جیما ہاور زندہ تہ رہ کنا ہو پھر ےکی دو علا ل کٹ ہوگا اور 
ا لکوؤ کرنا L8‏ کوک ا کی موت ن کےعلاوہ دور ے بب ا ہے اوروہ سیب ے مقدم ے٤‏ اا ر 25 اش 
راے ہی سک ارچ ویر ہک یات یہہ وکردوڈ کردہ جافور سے زیادہ زندورہ کے ہوں نے زز کرت می ہوگا اور ؤل ے ان 
سعط تآ ےک کن اکر اس ےک یکم زندگی باقی ہو رذن کنا بےےسودہوگا اوران شس مل ںآ ےکی یوک اس ےکم جو 
حیات ہے دہ جات خی ہے اور ابا تم یا کے بیہاں حیات خف کا کو انقباریں ہے کبوللہ یہ چاو رکا ب اورا کپ 
کک 


اذہ اھ وھ سے 


ته حه لم بو گلء ته صَار ر في کم افدر عَليهء 


ر آاب سکسموچھر O‏ 
ران گان يکنه ذب اکر لن لی لم نتر داہء ہے یٹ وَان ان درگ فداه حل 
لان ِن گات فيه ياه مُنْعَِرَ هند ابي حَيبة مايه انه البح على مَاذَگرتاه وقد وُجةہ 
ا لایختا ج إلى الّبّح. 
تھی : وراک شکاری نے شک رکو الا لیکن اسے کاڈ اکس اب اکر اتا وت تھا کہ اکر خا ری شکارک پڑت تو اس کے لیے ذ کڈ 
مان ہوح تو وہ کار ںکھایا جا ۓگا و9 یش ہوگیا اور اکر ا کون کنا غار ی کے لیکن نہ موتا تو سے 
کھایا جا ےگا ہوک اراک سے عا ہیں ہوا ادرف رت گی اڈ کچھ یں پا یگئی اور گر ھا ری نے کا رکو کرو کروی تو 
وہای کے لی عطال ہے اس لیے گرا رم حیات متقر بھی امام م ویو کے یہاں ا کی ذکات ذ ہے جلی اکم نے 
میا کیاادر فن پایاگیا سے ج بک کرات صا یں کی کے یہاں ڈن روات ت یں ے۔ 
اللغاث: 

اف که پ4 ا لک چالیا - ا مکنڈ اس کے کن ہوتا ۔ الید 4 دض طتمکن در ہونا۔ 
ارا تاوقت ہوک ڈ :کر کل ور ضروری ہوگا: 

مورت لہ ہے س ےک اکر شکارکی نے شکارکو پالیا لین اس ےچک اپنے قیخضہمی میس لیا ذ اکر پا نے کے بحدشکارکی موت یش 
اتماوقت با تھ اک شکاریی ا سے چ کر ذ کر لیا تق اس شکا ررکھان ملا یں ے »یوت فن کے بتر وقت با ہو ےکی وجہ سے 
ںار تکار لو گی تہ رت عاصل موی ے اورااس کےیتن میس ذکاتت اتارک خابت موی ے ایدو ڈ کے وہ شکار 
علا لیس ہوگاء اں اکر لیے کے بع دا تاوت نہ ہک کا رک وپ کر اے فر کیا جا کنا ہو اس عصورت ٹیل ذکیات اشطراری سے ہی 
ا لکی علت ثابت ہوگی اور ای سے شکا رکا کھانا مطل ہوجا ےک یوی کش مل ےکی وج سے اس بر شکار یکا جب ض نل ہوااور جب . 
ضا بت کی ہوا تفر رتپ ال کا کی وت یں ہواء ای لیذ افیا ریک ی ضرور ی یں ہوا 

وإن اد رک الخ ا کا ال ہے ےک اکرشکاریی نے شکارک کر اے زج کروی تو امام صاحب رای اورصا تین متا 
سب کے ہاں اک اکھاناعلال 2 ھ2 کے مال زع کے !فہک ذکات اقطراری سے می ملت ۲ یی یازن ٠‏ 
کے بعد رجہ اوی عل کا وت ہوگا اور امام صاحب ٹیڈ کے یہاں اس میں اکر رای تکار یں حیا تع یتر چوک فنع کی وج 
سے وو حیات نتم ہوچجگی ےا لیے ان کے مہا بھی اس کا رکوکھانا علال ہوک _ 
وڏا أرْسَل كله علي صَيْدٍ وَاَحَدٌ عير حل رقال مالك ايه حل ن خد بغي رسال اذ الارْسّال 
محص بالمَشار اليه ولا اه رط عير مء ن مَقَصُودَه عَصُوْل الضَیْدِ دا لا َقَدر على الوَقاء به اد له ' 
مك تله على وجو ماحد ماه فُسَقط رعارة. 


ترزچه: اور جب غکارک نے اپے (سدحاۓ ہے ) ک ےکوی غکار پےچھوڈ اور ای نے دوسراشکا رپ لیا و ہلال چ ابام 


9 ہے بر ات SAE‏ اکا م غار کے بیان س ۲ 
الک وی ف رات می سک علا ل کل ہے کیوکہ کے نے ارال کے خی ربا ہے کیوکلہ ارسال مشارالیہ کے سساتھ خاش سے نامھار 
نل یک شرف خی رمفید ے کین شارییکامتصدشگا ہل کنا سے کنا اس شر کو پور ار نے قاد یں ے یوک کت کو 
ا رنیم دیک یں ےک ےم رک ی نکرے دوایکوچڑےا این کااتار ماق موی" 
اللغاث: 
وا رسل پچ کنیا ءکھوڑا۔ او فاء بی پر راکرنا۔ اعیدۂ نس سکواس نے ی نکیاے۔ 
شکاری انور کے بر فکو مان ںیک 

ورت لہ ےس ےک ہاگ ری شا ری نے کک تکوکھا اور سد اک ری نین شکار کہا اور کے نے اس شکار کے ملاو مکو 
دوس راشکارکرلیا نے مار ے بیہاں دو دوسرا شا رعلا ل اور چا تد ے اما شانتی وٹ اورامام ا ول بھی اہی کے تاک ہی ںین امام ما کک 
لھڈ کے یہاں دوس اشکارعلا کیل ہے امام ما کک وٹ کی وکل ہے س ےک ارسمال مشار لی کے اتش پہوتا سے اور صو رر ست 
یش کے نے مشار الیہ کے علاوہ د ورا شکارکیاہے جو بدون ارال کے ہے اس لیے دوعلا یئوس ہوگا۔ 

ہکادکی وکل ہے سک ارال سے ین شکا رک وپ ےکی شرط لکنا ےکر ہے شا میشرط مالک کن مل مفیرےاوردی ٠‏ 
AE‏ یش ءکیونکہ مان کک مقصدشکار ہے خواہ وہ ین ہو با تیر ین اورک کو اس طر حک یلیم وک یں ےک م تم 
مرف پرن یکا شا رک نا ای کے علاو م کی اور چاو رک )اپا جب بیش راس کک یکن می مفیننیس ےت لخو موی اور ا کا 
کول اتپا رکد ٢وک‏ او کا جویھی شکا رک ےگا وو علال ہوگابش ہشکر کول الم ہو | 


یس و رجح کت 


9 مرخ د 


لن بح ية یق بالزْسَال على ا وَلهذّا تشترط السمِيَة عند ورالفغل واحد 1 و 


ادر 


بخلاف چ الشائین سمي 3 واحدق, لن الثاني تصیرٌ مبوة بفعلي غير وء ابد من ن¿ تسميَة 
ری تی لو اَسْجَع اما رق الاخرای وهُا مرو واد تاکن ب بتَسمیة وَاحدَة. 

تنجہ : اور اگمر کار نے بہت سے شکاروں پر کو روان ہکیا اور اوقت ارال ایک مضہ پڑھا اکر کے ب 
کومارڈ الات سب ای ایک تی سے علال ہوچا ین سے وہ رسال سے زع وا ہو جاتا ےجا کہم یا نک کے ہیں ای لے 
اوقت ارسال می شط ہے اول ایک ہےء اذا الیک تعیب ا ےکاٹی ہوگاء برخلاف ایک تعمبہ سے دوکر لو ںکوڈ کرم ال یل ےک 
ووسر یجمری ا نے حل ے مات مو جو لے کے علاوہ ےہٰذا دوسربی تن ضروری ہے یہاں ی کک اگ ری نے ایی جکر یکو 
درک ری کے اد پر رک اور ایی مج ان دوفو ںکو کردا و دنو کر یاں ایک نمی ے صا ہو جا 022 

اللغاث: 

اسم ی نام لیاءمرادکمیر ڑھی۔ و مز ة4 ایک یا شا ۃ ہکرت اض جع پل ٹیا۔ 


7 022 جلر(م) رووا e‏ اکا م فار کے یا مل € 


1 اک مم ایر ے متعررڈکارعلال ہو ےکا 
صو رر ستل یہ ےک اکر شک رگی نے ایک مرج یہہ ھکاس ک تکومتحددشکار روا کیا اور کے نے ایک نی دوڑ 
س سب کا کاء تام کروی تز ی ایک تی سے تام شکارعلالی اور چات ہوں سے یوک باقتت رما لیے پڑھنا زج کے و ہی 
پڑ نے کے تقائم مقام سے اک لیے بوتت ارال یی شرط ءاور ای یکل کے یی ایک تی ت ےکا ے اورصورت ستل یں چوک 
س ایک تی ے اس لیے ایک کی ارال س بک عات کے کان ہوگا اور ای ایک تہ سے سارے شکارعلال ہو جا میں گے۔ 
ن ا اک الک د کا ان بین کے می غا مول أو و وفری 
تام موی رہ یہاں ل سی ذ کر نا تحرو ےلپ زا ملست کے لیے مود ضس بھی ضروری ہوگا اور چو سے میں تح روک ے ای 
ل دور ی کرک علا یں موی ہاں ارتل ایک وشلا کی نے اوی یی جک کے دوکر یو ںکولٹای اور ایک تی وار ے دولو کو 
کیا تو ا سے ے دوفو بر یاں علال ہو ںی > برک ج لن میں ند وی ت پھر تمہ می ںبھی ھر وی ہوگا۔ 
EOE TEEEFEEEEFEEEE‏ 
کے ليقع لرْسَالء رگا لكلب ذا اتاد عَادَته. 
مم : ج سن نے بج کو( غار کے لے ) روا نیا اورشکار پر قادو نے کے لیے لے تےکھات انی پچ رکا رکو پک راسے 
7 کوک نے اہن ا کی طرف سے فا رکی تیر ےہ استراح یں ہےء رارسا لکشتم ہیں 
کر ےگا اورا ےی کے کم ہے جب اس نے جج کی عادت افیا رک ری ہو۔ 
اللاث: 
نھد( چج۔ کن پمپ گا ہکات گی یکت ر حبلا پال قیر۔ (صید) ۵ 
ٹاسٹر احة ۲ رامیل ۔ اعتاد ) عات ڈال لطر ذاختا رک ی 
کار پا نے میں حا خر م: 
ورت ستل یر ےک اگ ریخ نے سکھاۓ اور ہد جائۓے لے عب ےکوشکار کے لیے روا کیا اور ج نے ای ارت 
کے مطابقی غا رک نے سے یع کات اکر شک رکی مد ہی رس کی اور پھر ضار ملک کے اسے مارڈالا ت2 ا کک کے لیے دہ شک رعلال 
اورمباع ہے یوت یہاں کیج نے جو وف کیا ہے وہ غا رک وچا ے کے لے ایک حیلہ ہے ءآرا مر نے کے لیے اس نے توف 
تی سکیا ےء اس لیے اس کے اس لوقف ے ارال شح یں موک اور وہ جب کا رک ےگا نو ا کا خا رعلا ل اور مباحں ہوگا۔ 
ای ط رح اک کوک کیاکی کات لگا نے کا عا دک ہوجاۓے اوراس کے خی روہ شکار ہی نکر ہو اسک بھی مھ یمم سے ین کر 
ایک آ د می کت نے اس طر عکی ترک کر کے شکا کیا ہواورکححات لگا نا ا لک عادت مہوت اس ط ر کر نے سے ارال تم 
جو جا گا ا؛ر ا لک ا کیا ہہواشکارعلا ل یں ہوگا_ 


(IL BERA ISE: الال‎ 3 


سے5 3ہ ر سے سے صر ابل ےبد ٤9ےے‏ 3 و س 
ا موی و لن الإرْسَال انم لم 


جا ہے ےئ ہے ۴ ہے 


تن چہ: او گر کے ہچ مارڈالا ےت ہے اور عکواس کے ما ایک نے ھوڑ ا 
تیا تو وولوں ششکارکھیاۓے ہا ہیں کے انس س ےک ارسال موجود سے اور ابھ یک تفع یں ہوا سے اور اس رع ےکرک نیس نے 
شک رک طرف تر یکا اورت رای شکارکواوردوسرے شکارکو جالگا۔ 
[اخذ) ب ور می( رر پیا سهم تر طذاصاب 4 جااگا۔ 

وقتہ کے اج رووشکاروں 071 

لورت سل ہے س ےک اکم شض نے شکار کے ے کے کو روا گیا اور کے نے ایک خا رپ کر اے مارڈالا اور یرد وم 
ڑا اور ےگھی بارال 5 گم ےسک دوٹوں شگاکھاے جا یں کے کیوکہ کے نے بغرتو قف کے دوٹوں غا رکیا سے اس لیے 
ارال باق ے اور بوقت ارسال جونشیہہ ہیی ووی بای ہےء اذا ایک می تعیب دوفوں کے ےکا ہوگا اوردونوں غار مزال 
ہوں گے جیےاک رس ننس نے شکار پر جم مارااوروہ تب دوشکا کو گااوردوفوں م گے دٹوں شگارعال ہوں کے ای طرحع مور تد 
سی ںی دونوں شکارعلال اور ج ئن جہوں گے_ 


رو ت ا سے سے مر پچ مھ و 


َو قل الول َم عليه طوياا من النهَار تم مر به صد ار قله لا یڑکل العاني ي لانقڪا ع الرمَال 
بمکیه ادا لم یکن ذلك حیلة للاخذء وَانْما گان استَرَاحة بخلافِ مَاتقَُم, 
رچه: اورا کے نے بے کا رکز کر نے کے بعددن کے لیے ج ےکک اس بر ڑاد ہا کرای کے پا کی سے دوس ا یکا رگ رااور 
کتے نے ا ےکی ارڈ الا دوسرا ھار سکھیا E E eA EE‏ 
کا ر بے کے لیے حیل کی س تھا ری آرا مک ن تھا برخلاف اس مورت کے جو بی گن ری ے۔ 
اللغاث: 
جنم پار نهار یدن لم رکز را۔ مکت شرا 

1 00 

صو رت ستل ین ےک اکر یکپ میم اور رصل نے ایک شکا رک مارڈالا ادردن کے بیشھت رج ےکک ای کے یا پاپ ر 
اس سکوی دوس یگ را اور کے نے اس ےبھی مارڈالا تو ا بم ىہ ےک دو سرا کار لکھایا جات ۓگا یرتک پیل تکار ےآ کے 
بعد کے کا اس کے پا مراد ہنا بلا دج ہتھا اور ال ہر ےکی وجہ سے ال ےکن بی ارال توت ہو کا سے اس ل کہ برعت شکار 


رافابط یربہر یںممججر ےی معاشس 
کے کے لیے یمیس تھا بللہ استراحت او رآرام کے لیے تھاء اس لیے اس نے ارسا کو شی کروی اور غی رٹ تل کے کا ھار 
ملا ل نیس ہےءاہپرادوسراشکارعلا یس ہوگا اس کے برغلاف اتل می جوصورت میا نک اگئی ہے اس میس یج اور کے شرن شاو 
استزاحت کے لیے تھا اورت یی اتا عو مل تھاء بک وہ شکارپگڑ ن ےکی نم ہیی ای لیے اس مف سے ارال شع یں ہوا تھا اور اس 
مورت ٹیل شکا رعلا ل تھا- 


اب 
ےم“ ا کی 


ولو أَرْسَلَ بازیه ۾ الْمَُلمْ عَلى صَيْدٍ قوقع على سىء د ثم اَم الصَيْة فَاحَذة وله انه ڑكُلء ء رھدا ادا لم 
یمکٹ رَمَانا طویلا لاسرا حة وَانَما مگ سَاعَة عة لكين لما باه في الب . 
تنجد: وو تد وت رو وس پچ اکر کے اسے 
ڑا اور مار ڈالا تو ود شکارکھایا جا ۓگ اور یراس صصورت ٹیش سے جب با زرا م کے کے لیے زریادہ دم یک تہ رکا ہو بل کات کے 
کے سے پر دیک کا ہو ء اس وسل کی وجرسے جے کے کے تلق ہم یا نکر کے ہیں۔ 
اللات: 
ل[بازی) تتاب مع لم معا ہا الم یکت 4 یبر ے۔ 

مول وتلل ے: 

عور رٹ متو پا لکل وا ےک اگ رسکھاتۓ ہوئے باز نے ارسای کے بع رحسب عادت پاھے وروق کی اورا کے بعد 
کا رکا اکر کے ا کا کا م تیا مکی تو کا رعلا لی اور چا م سے > کیو با زک فط رت بی کی س ےک وہ بد واو ق فکرتا ے اور نشان وظیرہ 
کے کے بعد یی م ہک رتا ہےہ ہال اکر می مدکی وق فکرنے کے بعداس نے ایی کیا تو کراس کا سکردہ شکار صلا نیس بہوگاء 
کیونکہزیادہ دم تک نے ق کر نے سے ارسال نف ع ہو جات ےگا اور انقطا رج ارال سے عل ہو انی ہے۔ 


>5 را کے ہ ےد رل ر یىی 2۴ س ے ورو لمك و رت 
ولو ن ازا معلا اخ صدا مل وک یری اَل انان آم لا یگل او لوقو ع الشاك فی الرَسَالِ ول 
سدو و 

- بْب الإباحَة بدونه. 


تنجچہ: اورکھاۓ ہوئے پا نے ششکا رکو کر اے مارڈالا اور ہے “لوم ہو کا کی انان نے ا ےچھوڑا سے ا یں :و شکار 
کی ںکھایا جات ۓگا یرتک ارال یٹس شیک واخ وگیا اود ہرون ارال ابا حت غات ہو لی - 
اللات : 

لایدر ی علوم نہ ہو۔ بإ باح ة4 علت, چا موتا 


ا موم ما کیک کے التو طا ری جانو رکا شکارکھانا: 
کت اور باز ویبرہ کے کے ہو ے خا رکی حل تکا دارو یدارم اور ارال بے ہے لئاجہاں دولوں یں یلم زان 


راب ARA SSE‏ ےمان ےہ 
مت ہوںگی وہالل طت کات ہی اور چہاں ہے دولوں ا ان شس لوی ایی ج محرو م ر ےکی وہال علت کا تمو یں ہوگا یی 
وج ےک اگر پاز ونیم رہ کے ارسسا کا ی او رچیف یعلم نہ ہواورارسال ٹس کیک ہو اک کی ہوا کا ر عل اور مہا الاستعا لال ہوگا_ 


ال وان عَتقَه الکلبُ وَلم بَجْرخۂ لم وگل ون اجرح رط على اهر الرْرَايَة على ارتا هدا 
ذلك لی اه جل پالگشرء وَعَن بی حَیْقة ودای اه ادا کسر عضرا قعل اباس هن جرح 
اة هي كالْجرَاحَة الكاهرةء وجه الول أن المعتر جرح ينتهص سب رلإنهار الم رَليَحْصل ذلك 
تنجد: فرماتے ہی ںک اکر کے نے خا رکال ھون لیکن ا سے نی سکیا روق رک لما ےا بو ا اہ را روا 
کے مطا رق شرط ہے جلی کہم اسے بیا نکر ہیں اور یر ضا حت ال سللل می ںآ پکی رہنمائ یکر ری س کک عضوو ) نو ڑنے 
سے غار علا ل یں ہوگا ‏ ححضرت امام اکم وای سے مر وی س کار کے نے شفکا رکاکوگی حون ڑ نے کے بعد اسے مارڈالا تو اے 
کھانے سکوی حر نیس سے ا سل کے بای ٹم ہے ءلہا ہا ہرئی نٹ مرح ہے۔ 

قول او لکی وکل ہہ ےکہ(حلت کے لیے ) ایا تر ے جوخون ہی ےکا سبب بن او رض وو ڑنے سے مہ بات حاصل 
ہیں ہی لہا کااکھو لے کے مشاہ وگیا۔ 
اللغاث: ۱ 
تق کاگوٹ۔ اکس ۰۸74 پک وظیرہ۔ وہ اخ زٹم۔ یتوص 4 صلاحیت کنا من انا نهار 
الدم خرن بانا۔ الخنیق پگ اگھوٹ کر بارت _ 
ک کو لے سے مرنے واس شکا رگم : 

صو رر متلہ ہے س ےک اکر کت نے کا رکا اکور کر ا سے مار ڈالا از کی کن نو وو شکا کی ںکھایا جا کے گا کیو 
شےکارکی ہلت کے لے ا سے ڑن کر نا حطرط ہے ےم ظا راردا ےکا ے اورصاح بکتاب ال = لے ولابد من الجرح فی ظاہر 
الروایة کےعنواان سے اسے باک یک رآ ہیں+اورامی شرط سے مہ پاک یکر یک ہار کے نے شیک رکاکوئی کضو رتو دی اورا 
کی دج سے شکا رع گیا تھی دہ شکار علا ل یں ہوگا »یوت نس رگ اکھو نے سز یکر حدم سے ای ظ ری شوو ڑ نے :3 
بھی حدم ہے۔ 

ال کے برخلاف امام ام ولٹھی سے ایک روابیت پروی ےک امہ کے نے شک رکاکوئی عضوتو ک را سے مارڈ الات اس شکا رک 
گیاناطال کے اوراں نکی تزع کی ے یوک کض ووتو ڑنا شک رکواندروٹی زم انا ے لہٰذا شس طرں ظاہری مکرنے سے 
شکارعلال ہو چات ہے ای ط رع پاضفی اوراندروثی زم کہ نے ےکی دو عطال ہو جات ےگا۔ 

وجه الاول الح ظاہرال روا اورٹول اول کی ت س ےک حلت صیر کے ایا ڑم کنا مج رے جس سے خون - 


راب Lr AERA DIOR‏ 
جاۓ او رحضووڑنے سے تون یں بہت اس لیے اس کل سے شکارعطا نیش ہوک او رکضواو ڑ ع کون یکر چا نو رکو مار نے کے مشاب 
سے او رگ اھون کر مار نے سے غا رحلا ل یں ہوا اپ راکضوتو کر مار نے سےبھی طلا نیل ہہوگا۔ 


یق جج وھ 


ال وان شارگه گب عير ملم أو لب موي و گب لم بنڈگر اسم اله ليه بريد یہ عَمَدا لم يول 


روو پیٹ r.‏ 


لما ریت في دي عدي کاک وله اجه جُتمَم المح وَالْمَحرم فلب جهة الْحَرمَة نضا او حيطا . 
ہما روي کی وی راکو ا یح ر ل وا ت رھ ا س ع ا ی 


ترچه: فرماۓ ہیں راگ رک سم کے ات کلپ خی مم شیک ہ وکیا کو یک تایا ایی اکتا ریک ہ وکیا ننس پ ایکا اع کیل 
ایا تھا ای سے امام قد ورک وٹ کی مراد س کت اق رکا نا ھ مکی لیا گیا تھا تو اس شکارکوکو ںکھایا جا ت ےگا ء ای د کی وج سے جو 
کم درت مرک وٹ یک میٹ مل جا نکر یچ یں :اراس ےک اور کا اتا موا ےلازا ازرو ےت با بر بیاے احقیاط 
یت یرت وا 


شکارکی کے کے ساتم دو اکتا ی چا کے نو شکار عم : 

مور مئل ہے ےک اکر شکارکی نے سکھا بڑھاکراپنے کک ےکوشکار کے لیے روا ہکیاچھ راس کے کے ساتحدشکار سکوی 
دو اک شیک ہوکی یم ف یں تایادہ وی کت تاب اہ کے اکا میس لی کی تھ توا مم ہے ےک اکردوفوں کے 
یکر کا رر ے ہی ںو شکارعطال اورا یں ہوگا > یوت حض رت ع ری کی عد مث ث کل صا ف طور ب پر راحت ب کہ ”وإن شارك 
کلبك کلب آخر فلاتاکل فانك سمیت علی کلبك ولم تسم علی کلب غیر ك“ ی اگ رتہارے کے کے ات مکو 
دو رکاش ریک ہوجاۓ فو اسے مم کیا کیو نے اپنے کے اح ھا ہےاوراپنے علادہ کے کے میں چڑھاےءاں 
. فرما کرای سے یہ بات صاف ہوک یکیکلپ خیرمعلم وخیر ہکا فارطا لاس ے_ 

اس مل ےک یی یل ىہ ےکہ یہاں علا ل اورترام دوفو کا جتان ے کیو کلپ ملک مکا شکارعلال ہے اورکلپ یکم یا 
کلپ بو یکاشکا رام ہے اورضاطہ ىہ کہ جب علال اورترامکا اا ہوتا ے لوچ ح مت ب یکوتر بی تی سے اور تحخرت این 
سور جاور سے م وو بعد یت کی مر وی سے ”مااجتمع الحلال والحرام إذا وغلب الحرام“ نی جب بھی علال وترام کا 
اجا موتا ےت رام ی الب د ہتا ےہ مسرتو نص ے تاق وس ود ترک ہے( ا سکو 
سچھوڑ ا واجب سے ) اورعلال جا ا ص00 


َو رَه عَليه لكلب الثاني وَلَم بَجْرَحْ مَعَه وَمَاتَ رج الول يكره اكل لو جود المَشَارَك في لحز 

ققدم في الْحَرح وَهٰذًا بخلافِ مَاإِذا رده e‏ عليه بنفے فيه خیث لایکره ن عل الْمَجوْيي 
و یاو ۶ے رے کے ر و ر 9 و 

یس من جنس مل الأب قا تحن عارك وح بين فغلي الگلیین جرد محال 

تنجد ےت ھا 

تو اک اماتا کرو سے» وک پل نے میں ما رک موچور ےک کر نے میں مشارکت معدوم سے اور ہے اس صصورت کے 

برخلاف سے جب خود بی نے غا رکو کے پرلوٹایا ہو چنا ئی ای سورت میں اک کرو ہیں ے یوک یری کان لف لکلب یښ 


9 ہے ہلر) ANSE LIDS‏ اکم غار کے مان ای 
سے یں ےلپ زامشا رکم قق ہیں موی الہتہ ووکتڑں کے نحلوں کے درمیان مشا ر کت و گی کیو پات مو جود ےد 
اللغاث: 

لیخ جات زکرنے وال گنی کا تقاضاککرنے والا۔ المح ر م را مکرنے والا۔ مال خد 4 یڑ ناء و بوچنا۔ 

ق 

دو ا لھا اکتا اکر زی تک ےلو کا رعلا ل کروم ے: 

مورت تہ ہے س ےک ج کنا کلپ میعلم کے ساتھ وش یک تھا اراس نے صصرف شکارکوچکڑ نے اورکھیرنے میں ش کم یکی اور ڑھی 
کے میں شرکم نی ںکیء ہش یکرنے اور مار کا دا کام پیل دالے کت نے اضجام دیا تو اس صورت میس شکا رکوکھ کرو 
ےوک الکن وج مشا رک موبتودے او رک وچ عدوم ےا ےر علال ہوگا اورت یرام بلک روو ہوگاء اس کے 
برغلا ف اکر کی وی ن کاپ مطل مکی طرف شکارکو با کا اور کے نے اسے زیکر کے مار دیا تز وہ شکارعلال اور میا ہوگاءجڑی اور 
سک کے ارک پا کے اورک رک رکد معل مکی طرف اس لوانے میں جوحلت اورکراہ کا فر ے وہ ای وچہے ےک کو ی انل 
کے کے کین سے یں ہےء اس لیے دونوں نعلوں میں ما رکت مودوم ہے اذا اس صورت می ششارعلال ہے اور کے حل 
چوک سے کے کیک سے ہے اس لیے ای صورت می کن مشا رک مو جوداو ہے لہا ا یمن وچک اتپا رک کے جم نے 


ال مورت می شک رکوگردوقر اردیا ے۔ 

ہد د رو لکت جو (ari‏ میا ینا 
َو لم رده لكلب الثاني عَلّى اذل شد لی الول حَتى اس عَلی الطَيْدِ َأحَده تله لاباس 
اہن قعل الاي ار في الگلپ الْمرْسَل ُن الطَيِْ حي إِژ5اد به طلا گان تک لفعلہ 7 لفعله نه بتاء 


E: 3‏ سو 


عَليه قلایصاف الخد الى الت 


TS‏ و سوي بوت 


ء بخلافی مادا گان رده عَلي لان لم صر تبھا قيضاف اليھِمَا . 

ترنجد: اود ارزو کے نے ارک بے کے نی لوٹ الکن وہ لے کت پردوڈ یڑا یہا ںیک ےک یری کا وہ شکار پر 
لا ووم وا اورا کے پلک فا رڈ ان ان ےکا کے ںوی رج ن ے» یوت دوسرے کت کل کلب مرسل می ار انداز ہوا ہے نہ 
کہ تکار یش کوت کلب نای کی وچ کلپ او لکی طلب می اضافہ ہوا ے لپا غاٹی کل اول کے مائع ہو چا ےک یرہ وہ ای 
ہی سے ای ا کا کی طرف شو بی لکیا جات ےگاء برخلاف ای ورت کے ج ب کلپ ماف نے شکارکوکلپ اول پرلوٹادیا 
ہو کیو وہای یں ہوا اذا چگڑ نےکودونو ںکی طرف فو بکیا جا ےگا۔ 
اللغاتث: 

الما مَس باہم اک جیا بدنا۔ طض تت ہوناء تی زی کے اتک مکرنا۔ فا ی اٹ ڈالناء خی رکچھوڑنا۔ 

زا اب افتعال سے زید سے“ ی دہ ۲وا ۔ و الع 4 ہنی ذ گی و اشعد ن ک٠‏ چ دوڑا۔ الم یصر 4 
ود ۱ 


و الب © ہچ صر سم جک رع عوسی 
اگ ری ور سے و وکا کی در جج می بھی ش یک نہ ہو ا یکا 1 

ورت تہ یہ ےک اگ رکا مم کے سات کلب تی یا کاب جائل چ نے میس ش رک نہ ہو بل عر کلپ چائل ششکار ر 
اوت کی طلب اورشکار کے میں 7 یآ ئیہو اواب ہام ی نے شکا رکا ہو اس فصورت میس عار 
علا ل اور چائز چ اوراس ےکھانے می ں کو یکراہت یا باح ت یں بوک مہا ں کلب جال نے جوک یکیا سے د وکلپ کم اور 
کلپ رک کی ڈا کک تی ود ہے اوراس کیٹ لکا ےکک یک ب ”م ی کے ساتھ خاک ہےء شکارم سکاب جائل کے اور 
کل ک کو نکی نیس ے بای میں تو اک کب معلم کیل ے٣‏ سے اورآ پک یا ےک تال ع لکول قیقت اورحشیت 
نیس ہو ای ورت ستل میں شکار کے چاو نے او لک رن ےکواصل لی کلپ تام اورکاب مرس کی ط رقمو ےکر کے ال 
اور چا تر تر اردیا چا ۓگا- 

بخلاف الخ ا کا ال ہی ےک اگ کلپ جال کروی رک او رای طرف سے دوڑ اک رکاپ ملک مکی طرف لوٹ دے اور 
کلپ معلم سے پلک ار ڈا سےا اس صورت مس شکا حا نیس ہدیا کہا ب کلپ چائل ایح یش ر ہا بک اکل م وکیا او رکاپ 
معلم کے سا جح شک کو کے میں ا سکی شک تق ہوئی ای لے فیا رکو رونو ںکی طرف مضو بکیا جا ےگا اورعد یٹ ع ری کے 
بء ”وان شارك الخ “کی و سے ششکارعلال اورمہاں ہیں ہوگا_ 


ود 9 


قال رادا ارش ل الم لا َزَجرۂ ريي قازر بزجرہ قباس لصیدہء وَالْمَرَادُ بالْجر الاغرَاء 
بالصِيًاح عَلیوء 4 بالات زجار إظهار اب الطَلْبٍء »وجه أن الْعْلَ يرقم بم هو قوق أو مله گمَا في نسخ 
الاي والزجر دون الارْسالء لگونه بنَاء عله 
ترنجد: e TT‏ 
کار ٹکو مر نیس ہے اور زج سے مراد کے پر جن کراسے الک رنا ے اورا جا شی کے کے روات ہونے سے ز یا دق طلب مراد 
اورا یکی مل ہل سے سے ہے چی اکآ وں کے کا یس می شاا سے اور زجرارسال 
8 ہے۔ 
اللات: 

ارس ل یہنا غار بر ہا روچ وڈ نا جر € ناء بکارنا۔ انر جر ) ہککار روات ون ءدوڑ بنا از جره 
ا ںکوڈاناء ا لو ہگایا إغراء یچ بھارن۔ ط(صیاح پچ چلانا تا 
یک !یم اصول ضابطہ: 

صودرت ملاک ضا پڑنی ساد دہ ےس کاو کی ھل اپے سے انل سے اپ ہبش ئل سے ت ہیکت 
کین اپنے سے اد لی اورک تر سے تم یں ہوا ء ای ضا لی ےکوذ من می ین امہ کر ے لای ان تی کر 
اج کوشکار کے یے روان نکیا اور را سے مک ری نے برک کت کیارپ لکارااو رتا ی چان کے ات شکار کے ج 


ر ابر DOR Le‏ سب ہجو r‏ 
پ گا 7 یہا ںک کک ای نے کا رکچ کر سے کرد یا عم ے س کے دہ شکارعلالی اور چا ہے اور اس ےکھانے کو ی کرام 
اح تی ہے »وئ سورت متلہمیں ارسالی سل مکی طرف ارز ی ل طرت سے اور 9 اورا ہے“ . 
کیوکہ زج ای پبینی ہے اور ضاولہ می ےکن اپے سے ادف ل سے پا ٹیس ہوا اس لیے سل مکاارسمال وی کے زج سے 
ایس مکی اورشکارکو پڑ نے می وی کے ز کول اش اور لیس ہوگا بنا شکارعلال اورمہاں ہوگا- 
ساح پ کاب نے صورت متلہییل جیا نکردہ ضا لی کو ای عیبر ےکی ایا ےک جس رح ق رآ نکی آیچوں میس کا 
محا لہ ے اور ایت کل سے پال یں ہو ؛کیون کم ایی ہوتا ے او رمل اون ہوتا ےا ی رح پرا ال ادف ےنالب ر ہا 
ہے اورا سے پال یں ہہوتا۔ 
ہے سو ےل ر2ج - و ۾ بے ےر عو ووے ° ٤ی‏ ٹور ودر ° 9ے ہن سو ٹوو ورل 
ولو مله مَجوسي فَرَجَرَهُ مسيم فَانَرَجر لم یڑ گلء لن الّْجر دون الارْسَالِء وَلِهَٰا لم تعب به شبْھَة 
الحرم قاوْلی ان ليت به الْجل» وکل مَنْ لا تجوز َكانه كلْمُردٍ وَلمحرم ررك اة اید في 
ر چہ: اوراک ری بجی نے ک جک وچھوڑااورمسل ران نے اے زج کیا او رکا ا کا جر ما کی تو شکار لکھایا جات ۓگ کیو 
زج ارسمالی ےکم ت ے اک لیے ےم تکاشب اب تکاس ہوتا ہراس ے علت تو بدرج“ اوی ٹاہ ت یش موی اور ہر ووت 
جن کی ذکات جا کل ے کے مرن رم اور رآ تی نر کفکرنے والا وہ ا سلسلے بیس ہج یکی طرح ے۔ 
اللغأاث: 0+0 
لإا رسال اذ کات صفائی زز کرنا۔ 
اگرارسال کو یکر ے اور ہکا ر لدان نے شکار ہا مرس : 
صورت ستل ہے س ےک یں ط رح مائٹل وا نے نے میں مسلرا نکا ا رسال وی کے زج سے پال یں ہوا اور شا رعطال تھاء 
اط ر ا و یکا ہواورزجرمسل ما ن کا ہوا یہا بھی اک شتی ارسمال الب رہ ےگا اور 
وہ ادن ن ز چ ے بال موک اور چوک جو یکا ارال حت یں ےہ اس لیے برکور کلپ مرک کا کار طلا لیس ہوگا۔ 
وکل الخ فرماتے ہہ ںکہ رو ہآ وی سکی زکات جائزنیں سے کے مرم حرم اور جان بو چ ےک رہ تر کک ےڈ 
کے والا وہ اگم می جو یکی طرع ے من جس ط رع وی کے ارال کے بح امان کے ز ج سے شکار علا ل نیش ہوتاء ای 
طرع ان ٹش سے ہرایگ کے ارسال کے بعر سلدان کے زج سے فارعلا ل کس ہوک اور کر اکا کی وسن ارسا ل مسلما نکا ہو 
اورزہجران ٹیش ےش یکا ہولو شکارعلال ہھگا- 


رد ہد ود وکر ررر 2ھ قش ب ٹر ہےر پا ہے پ دے رر گے ےج و دے رر مر 2 پا 2 
وإن لم يرسله احد فرجره مسلم فائزجر فامد الصیذ فلاباس باكلهء لان الزجر معل الانفلاتِء لانة إن 
سقي سذ ور ي 3 


ا رووس دوروو روع ي اول فور ب وعرر ار مر ۶ 
کان دونة من خیث أنه بناء عليه فهو فَوَقَه من خیث انه فعل المكلفض فاستريا قَصَلَح ناسخا. 


ALES FARE STEROL dH $‏ 
تزچه: اوراگ کی نے کج کا ارس نی کیا اور ایک سلیان نے اسے زج کیا او ہکن ا یکا ج ہبج ےکر غکا ر پیز لای تز ا ےکی کے 
مکو کال سے »یوگ ز جا زخو وچو ٹ کی طرح سے »کوت ہراس حیثیت سے ز انفلا ت ےکم س ےک دہ ای پینی چا 
ال ہشیت سے اس سے بصا ہوا ےک وو مکل فک ھل ےل پنرادفوں برا ہو گے ای لیے زر شرا ت کے لیے نا من ہا ےگا۔ 
اللَات: ۱ 
طڑالانفالات پچ نکلنا موا 
ےکی روائگی صرف ملا نکی ہنگار کے با عث مول ان کا 0 

شاب کے تت مہ بات آہچگی س شل اہۓے برابراو جھئصل ےکی ضورع اورم ہوا تا ہے اس عبارت شس ا کو یان 
کی ایا ےج سکینفیل ىہ ےکا ری نے کے کا ارسالک کیا ء کک ا زخو دکاشکار کے لیے روات ہوا اورپ سی لدان نے اسے 
زجمرکیااورال کے زج کی وچ ےکتا شکار پ جھجپٹ ڑا اورک رک کے لن ےآیافذ ا یکا شا رعلا ل اود چا تر ےرگ یہاں بر اور' 
لقن تن ازخود سی کا شکار کے لیے روات موا رونوں چ ہے ہیں ادرایک ایک اعتپا ر ے دونوں | تی اورارفی ل اضر ت 
اس انار سے اع ےک وہ اگل ے اور ز جر اس ہنی ہے لپنرا اس حیٹیت سے زجراغدات سے ادن سے کان چوک زجرمکلف اور 
ملا نکال ہے اس اعقبار سے وہ قلات ے ایل ےلپ از جاور الغلا ت دوفو ایک دوسرے کے مراب ہیں+ اس لیے زج سے 
اغلا شورع ہوجا ےگ ؛کیوکہ اک سے مو خر ہے اور خرمقدیم کے لیے نار ہوتا یا ے۔ 


رد گے دورو رر ے5 و ہ کہوے سے ےو 


ور رل لِم گل لی ص وسمی فاذرگۂ صرب رَد م صرب قعل اکل رگد ِا رل گل 
وة أحَذهُما ف قله الاحر کل لان الماع ن الجر ح بعد اجرح لَایَخل تحت التغليم قحل عفرا . 
تھے : اوراگ لدان نے شکار پراپنا کنا چھوڑااور یہہ ڑ ھا اور کے نے خاک راڈ اور اے مارکرسس کروی چک راسے مادم 
کروی و ا ےکھایا جا ےگا اورا ہے نی جب دوکنذ کا ارما کیا اوران یں ے ایک نے فا رکوس تکمردیا چھردوسرے نے اسے مار ڈالا 
تو شکارکرکھایا جا ۓگاءکیونگڈش یکر نے کے بد کے سے رک نالیم ےت راف ل کی موتا ای لیے اسے معا ف قراردے دیاگیا۔ 
انریا 4 برابر ودنا ہپس ہوناء ایک یکم یا درج کنا سی 4 نام لیام اللدپڑھنا۔ وقد س تکرناءلاخرکرنا۔ 
صورت صلی 

مور ستل ہے ےک ہاگ سی ملمان نے نے گے ہے پڑ کر اسے فار کے روا دک اور گے نے شا روپ کر اے 
با ہکرس کرو ی نچ رددپار عم کر کے اے مارڈ الا ری ے دوکؤں ری پڑ کر ہیں فار کے لے روا گیا اوران مل سے 
ایک نے نشکا رکو مارکرسس کیا اور دوسرے کے نے شا رکو مارڈ الا تو ان وولوں صورتڑں یں شکار صلا ل اور جا کر ےوک ایک رجہ 
اراو یکر نے کے بح دا ےڑک کرم کم کے تت داق ل یس سے اس ھک جکواس طرںح کیتعلیم و کن ی ہیں 


ج ORE DIORA i‏ عععاشس 
س کرو چاو رکوڑ یک نے کے بعلدڑک جاے اور با کک کےآ ےکا ظا رک ےپ اکا کرس تکرنے کے بعد ککت کے نر ک عےکوینر 
قراردیا جات ےگا اورا ی کی اس ترک تکومحاف قر ارو بی گےء اور ہے ایا ہوگا کے ای نے ایک بی لے اورایک وار یش خا رکو یکی ہو 
اور تلا ہر ےکم ایک بی لہ سے شلکا رک یکر ےکی سورت می کا رعلال ر پتا ہے اس لیے اس سورت سی شکارعلال ہوگا_ 


رہد ۶5ہ سے ہی کر IS‏ سج ٹر رھ سے ۔ رہ i‏ ے ڈ ں٠2‏ لگ کم ت6 
ولو ارْسَل رجلان کل واج مهما گل قوق أحَدهُما وَقنَل ار أل ما ل والملك للارلء لان 
الأول أَحْرَجَه عَنْ خٍَ الصيديّة إلا أن الإرْسَالَ مِنَ الثاني حَصَل عَلی الصَیْدِہ والمعيرٌ في ل 


ر 


وَالْحِرَمَة حَالَة لاسا لم يحرم بخلاف ما اذا كان الإرسال من الثاني بَعْد ےت سے لصید 


بجح اگل الأرّل. ۳ 7 

تیجد 7 ھت سے سم سس0 ا اور د در ے نے 
اس کردا ت2 شکارکھایا جا گا اس دی کی و سے جو ہم نے ہیا نکیا او لیت پی کی گی ؛کیوکہ پل ی کے نے ششک کو 
مرت کی رت فان کے گر ا ی حون رت ات رت مکی ا 
ہے ہداشک رما مکی ہوگاء برخلاف ای صعصورت کے جب د ور ےکا ارسا لکلب اول کے دی کین ےک وجرے خڅ ر کےصیریت 
سے کے کے بعر ہوا ہو ٠‏ 
رئاف ہز یں و س 

مورت مل ہے ےک اکر دو الگ لک آ دیول نے اپے اپ کے تھے پ دک ریس شگار کے لے روا کی اوران م 
606 سو پلک اسے س تکردیااودد کے کے کے نے اک کا م تما م کروی تو ا سورت می کی پرکورہ شکار 
سس سی پیل کے کاک ا یم کک نس رر ری یس 
فور ارو یں کے اورشکارعلال ہوگا_ ۱ : 

والملك الخ رس س ےھ ھا اھ سر اھ 
فو وت رن رات ا لے اق کے کر ات 
شکارنشں لی علال ہوگا یوک دوسرے کت کا رسا ل کی اک وقت ہوا تھا جب شک رکی تید ہت بای تی ء ہیا نک بات س ےک دو کا 
کی کے زی ہونے کے بح د اک کے پاک پا بوادر چون عات ررمت کی مال ارسمال بی کا انار ہے اورکلپ خان کے ارسال 
کے وقت فکار کا رتنا ای لے اس کے مار نے سے شکارعلال موک اورا می قرمس کش ROL‏ 

.ان اگ دوس رۓٹھس نے پیل کے کے سادا کے کا ارال کیا ہو بک پل کتے کے کوٹ یک سے اورصیدی تک 
0 این و ری ا ت می کلپ خان کے وار سے مر نے دالا ہی شار علا لکل ہوگا ینہ اس تصورت 
کلب انی کا امال شکار ری ہوا ے٠‏ برک چاٹور ہوا ہے ادرعلت کے لے ارسال علی الصی دک اتتہار ےہک 
ارسال على المجروح کا “ 


RAE SARL DIOL Hg 


ال یں ہے با یکی س ےک کاب لصید ووضلوں رشقل ہے جن میس ےکی ل حیوانات سے فا ہک نے کے بیان 
ٹس سے اورووسری آل جمادات سے شکارکرنے کے سلس میں سے اور چون جیدانا یکو جمادات بذ قیت حاصل ہے اوران شل روح 
مو ے یز ا کال اختیاری ہوا ے اس لیے اتات سے شک رکر نے کے احا م وسا لکوجشادات سے شک کر نے کے اکم 
سے بے میا نک یا گیا ے۔( عا ) 


ج ہر ٤و‏ ا وے ےٹو ٤دےر‏ تج اہ 


وَمَن س سَمع جسا نه جس صَیْدفَرَمَاه او َرسّل گلا أو بازیا عَليه فَأصَابَ صَيدا تم تبن انه جس صد حل 


وے ت 


نت ای مار کال قق انید ونای عق لی بن ود لیرز او 
الحرم او تی ان لت َ تبت الإباحة في سىء م ف لاف الا ع نه يور في جلرخاء وزفر ماي 


حص مِنھَا ماو كل لَحمهء ن الارْسَال فيه ليس لأإباحة. 

تڑچہ: ج ےرل 1ہ کک اورا ےا رکآ ٹب ھک ای پر تی مار با اس بر کے یاب زکوروا کیا اور تیر کی شک راو پاک 
چرسیر دا ہواکہ وہ شا رکآ ہریت جوشگار ات ھآیا ے دوعلالی ے نواء و ءکوئ بھی کا رہ کیک اتی نے فک رک ےکا ارادہ 
کیا ے٠‏ شرت امام الو لوست وای سے مرو س ےک ہاھوں نے ال سے فز ےکنا کیا ے؛کیونکہ ال لکی حم تخت ہے کیا کھت 
تی ںک فز ےکس یبھی جے میس اباحت اب نیس مون ء برخلاف درندوں کے ؛کیونکہ اصطیادا نک یکھوال می اش انراز موتا ےء اور 
ام ذف لیے ا عم سے یر کول اعم چانورو ںکوخمائ کیا ہے ؛کیوکہران یش ارال اباحت کے لی ےکی ہہوتا۔ 
اللات: ۱ : 

جس ٦‏ ٹکٹ پٹ ر می چ تی راندازیکرناء پلا یٰ0 
شا رن ۔ طط حت ہوناء شی ہوا E‏ 


اکر شکار کے کان ے تیر مارا موت شکارعلال 
ور رت ستل بی ےک اکر ٹا شکا رک یآ ہٹ اورا وا ڑ کی کرای نے تیر ماردیاء الآ ٢ٹ‏ پا بے ۰ 


1( الم جلرزم) NSS RDG‏ اجام شار کے میا ناش ۲ 
سدجاۓ ہے کے اور پا زکوروا کردا اورایک ششکار پات رک گی تو ا سکی صلی کے تل کیا عم ہے؟ اس سکس میس ا پرا ردان کا 
فیصلہ ہے س ےک ہاگ تیرای مانو رکوک ہین سکی شکاربی ےآ فک یی تو وہ انو راگ ماکول الم ہوگا تو میا الائل ہوگا او اگ تمر 
)کول لم ہوگا تو ا سک یکھال وغیبرہ میں عات ایت ہوگی ءامام ابو رسف لف اتے ہی ںک اکر شکارکی نے غ زی آم تک نکرتیر 
انرازگ کی اور پھر دو تی شکارکو گا تو شکار علا ل کد ہوگا اوگ خرس این ہے اورا ےکس بھی رت اما نت کن 
۱ ہے اس ف ےکآ مث پ ہکیاجانے دالا شکار ملا ل کیل ہوگا۔ 
اس کے برخلاف اگ رآ کی ورن ےکی ہو اور چک سی پاکول الم شکارکونک چا سے تو ا کاکھانا ماج موک کیرک کار 

کے سے درنر ےک یکھال مل طہارت پیا مو لزا درند ےکآ مم ٹک نکراک تی چلا گیا اور تیردوسرے کول امم شکار جا 
گا تو ای شی عحلت پرا ہو جاۓ گی 

ا وزفر شير الخ فرمات ہی ںکدامام زف رٹ کے یہاں اگرشکاری ن سی غیر 1 کول !اعم چانو ر یآ ب ٹہ نکرتیرانداز یکی 
اور تیر کول عم جا نو رکوڈگا تو ا سکیاکھانا علا نیس ہے کیک خی اکول پیم چا پوروں یش ری اورارسال ا نکی علت اوراباحت 
کے یس بوت اس لیے ا نکی ہ ٹک نکر تیر ماراہوا شکا رعلا لک ہوگا چئ رکوہ اکول اکم ہو۔ 


وو مت یی و اق ودای یر ای او PSE‏ و یس و COI‏ رہ 
وجه اله أن اسم اليا يحص لماكل رامعل إِصيلبادا وهو فمل ماح في تفم اة 
لاو ترجع الى لکل بُ بقذر مايقل لحا وجلا وَقَذْلَتَِّتُ إا لم يقل رادا وَقَمَ اصَطيَادًا 
صَاز انه ر مي إلى صد فأضَابَ عَرَة . 


نگم : اہ رار وا کی دم ہے سکاف اصیاد )کول ام کے سات خا اکٹ ےپ الل اصطیاد وع ہوا اور یل نے 
اح ہے او رکا ےکی اباخ لکی طرف راع مون ہے ء اہن اک مق د ارہ ا حت ثابت ہہوگی ج مقت دار یگل بو لک ے۔خراہ 
دہشت می ہو کال ممل اور یکی حت ٤ہیں‏ ہوٹی چ گل ہے قو لی ںکرتاہے اور چ شل اسیا روات ہوا ت ایا 
وک گی اک کار ی ےکی شکا شأکارکی طرف تیرانداز یکی ادرتردوسرے شکارکو جاک 


اللغاث: 


الاصطیاد ) ارکرن کول کات انے دہ پور کڑھا کشر نے ات دی چ 
الاو ل ال کنا لینا کھاتا۔ . 
ا ہرالر دای کسی تو چی: 

صاب 20 ھ2۰۰ وکل میان ہے چنا نجرفرماتے ہیں کہظاہرالردایمیش جوم لی 
شک رکوعلا لی قراردیا ےو ای سے ممازی مرا دش کی ملت یں ےکی کاردا ما ام ہے ورن ی کول الھم ےک 
تار مراد نیہ ہب ےکم جس شکار یس جس در ہب ےکی علت ثابت موق ہے دہ غبت موی چناچہماکول لم شکار میس بی عل کوش 


۶2 الیل (ULES BEGE ESOL!‏ 
لوست سب مل مو ہوگی اور س بکوعلا لک ےکی یمر اکول الم کے پوس تکوعلا لک ےکی اور قز ویر س بیس ملا 
ہر اتان کے ضر سے ی اور با ےکا فصو وضرورما اک ہوا مم 

ایل کی ضردرت اس لے بی لآئی ےک ات امیا وتن کا کر مرف کول الم کے اتی نا یں ےک گر 
کول عم جانور تر اما اص ان ضط اش کر کک ایک عاملفظ ے جھ رکا پر صاد ںآ ہے لڑنی جہا بھی عار پر 
رافک گی ان لیا اط ناخ دشار کول الم ہو ی یر )کول العم ہواور چوک اصلیا نل مباح ے اس لیے وو 
ہرعائل یل مسا رہےگا۔ ۱ 

را سکرس شکا رک اپاج کا صے ماراگیا ےا ا کی تفیل تو ہم نے بیان ہ یکروک س ےک اکر پاکول الم ہوگا تو اک 

گوشت لوست سب علال ہوگا او راک رخ زمر کے مال و تیر کول مم شکار ہوگا مشلا شی راو پھیٹریا وی وت ا سک یکھالی میں علت اور 
اا حت ثابت موی او راگ رش رہوگ ن کی کی شس لت واباح یک جو نیس موک ؛کیونک فز رس تین سے اورا کا لگوشت 
ست یبھی چ ڑ میں عل تکوقو لا سکرتاءصاحب پرا نے وقد لاتبت الخ ےا کل یا نکیاے۔ 

واذا وقع اصطيادا الخ فر سے جک ماس کا مآپ بک اگرشاد بے تارا زی ہوئی از دوفاندے سے فال کم 
موک واں یں ملت ابت موی پھر ای کے ضرر ےنا شت موی ءا یکی مال لول سک بیش کیہ شکار ر تراندازی 
00201 یراک کے علاد ہ دوسرے شکا رکو جا لگا فو اب دوسرے ششکار کے صب مالا می اخم چارئی ہوں کےا رر صورت 
یلرل گی صاب اورشکار کے شب حال ااا کا ابراءاورنفاز ہوگا۔ 


د ا و O,‏ وے ہد ے 


وان تبین ا سے أو خیوان ن هلي يحل الْفضَاصبٌء لان الْفعُلْ لیس باصطيادء الط الداجن الذي 
اوي الوت ا لی ء و گا اي الوق بمنز ليه لابا .. 

رچه: اوراگر بے ظاہ ہوا وو( آ ٹم یآدی پات ان رک٦‏ ہی تو کسگڑاہواشکارعلا لس ہوگاءاس ل کنل اصلیاد 
ٹین ے اوروہ مالوس رنه وات رون سر تا ےوہ پال ے اور پا ہرانء التو ند ےکاطر کے انل وکلک وج وچہے 


تو نے مان لات 

للقَات: ۱ 
الا جن یہ پا اه کرد ای ۸4ا: ت,گرناءرہناءآ چانا ۔ طالیٰ 4 برن۔ و ندم جوا 

مل اموا 

ارآ بث نمر رک ہوق رماش بیا: 


مر ےر ےج CUES ES A E‏ 
گیل اور اتو انو کی ہواور ا ںآ ٹکو نکر 7 انرازگ ہکرنے س ےکوی شکار مہا سے تو وہ علا لآ ہوگا کبولہ یہاں جو تیر 


راب AE SPREAD‏ 
انراز ی یی ے وہ اصطیادگیں ےء عالاتگ حلت صیر کے لے سب ے بلک اصطہار ہونا ضرورئی کن و 
اصطیا یں ہےاس لے ابتداء ی ہے عل تک نام ونان م گیا اراب حم تکاصفایا مکی _ 
جل اور اتو مانور: 
ک رے و و 

والطیر الخ مات ہی ںکہ دہ مانوس پرندہ جود نگھر اوھ را ررر تا ےکن را تکوگھروں میں چلا تا ہے باد رل کے 
یڑ ی وقیرہ ڈا لک اہی اور پا تو بنالیا جانا وہ سب ید ہو نے سے ار ہو جاتے ہیں ادرا نکی آ مہ ٹک نک ضا کر نے ےکی 
ماب شل علش پرا موی یوک تل اصطیا ٹیس ے اورعلت واباحت کے لیک اصطہارہوزا صروری ہے۔ 


و ر ٴ8 و ٤و‏ دھوے دج 


ولو رمي إلى طازر َصَابَ صَیْدا ومر ابر ولایڈری وَحشِي هو او عير وشي حل الصَيْد ن ار 
اوځ ولو رمي إلى بر ااب صدا يدري َه م لہ ليجل اَي الضل ف سياس . 
رچه: اوراگر شاری نے بن ےک طرف تیر چیک اوروہ دوسرے شک کو جا گا اور تہ أُڑگیا اور ہے بات معلوم یں ل 
وہ برندو وس تھا باقیر وة شکارعطال موک کوت پندے یں وی ہوا خظاہرےەاو راگ شکار نے اون کی طرف تر ھا اوروم 
کی شکارکون کیا اور معلوم نہ ہو کا کوب دکا ہوا سے ا یں لو خا رطا ل نیش ہوا ال لی ےکہاوٹف شی منوس ہونااص٥ل‏ ے۔ 
لائر ہبی ر خی ی الو ی کی ہوناء فی ہوناء خی منوس ہوا انا ) پرکا ہوا اوف. 
بھاگا ہوا وٹ ا الاستیتاس ‏ مانول ہوناء متا سبت رکھنا_ 
اکل برف کے شکار ہو نے با نہ ہے سی ایل 

صورت لہ ہے س ےک ضار نے ایک رنہ دعا اور ای پت چلادیا لین تر جا کی دہ برندہ گیا و 
اتو ا سکی دوصوریں ہیں _ 

۱ (ا) دہ دہ وی ہواور ا کا وی ہون معلوم موتو تکار لال ے» اک طم اکر ا کا وش پاغیر وی ہو معلوم نہ ہون بھی 
کا رلا ل ے :ہوک پرندوں میں وی ہونا اصل سے ہنا مکواس کی اص لک طرف بتر دیا جا ےگا اورا سکی اصل حال یکو و بت 
ہوۓ اس یوی ہو ےکا گم کا یں کے اورا کی ج جو شکار مار ایا سے وو عطال ہوگا اور اکر وہ برندہ پا لتو اور ای موتو شکارعلال 
نیس ہوگا اور گر 2 بارا اورو تیراونٹف کے علا و و کی ششک رکوک تو ا سک یبھی ووکلیں ہیں _ 

(۳ )اکر اوشف 1 بہو یا ا ںکا گی وروی ہوا معلوم نہ پوو ان روتوں صوراوں شس شا رطا ل یں موک کوک اوف کے 
لی ہونے بای کے کی اور اعم ت ہون ےکی ورت یں اسے ا کی سی ا یکی طرف شف سکیا ےکا اورا یکی می 
الت چوک اسحیناس اور ای ہو ےکی سے اس ےا یکی طرف ترانداز یکر نے می تل اصطیا وکت نہیں ہوک اور جب کل 
اصطیا ویش موک تو کا رملا ل جج ینیل ہوگا_ 


ر (ALS ARA YES i‏ 
(۳) اور اگ ر اوت کا رکا ہوا ہو ونا معلوم ہواور ال کے وی ہو ن ےکا لقان ہونذ اس صورت میس شکار صلال موا کیو 
عالت کے بد لے سے اکا مکی بد لئے سے یں ۔ 


ت کے ر9 ٌُ 


ولو رى إلى 8 اوجَرَا٥َق‏ قَاصَابَ صَيْدًا يحل في روايَة عن بي يوسف مااي 
آخرای نه لاحل ل اة يها . 
تنجدہ : اوراگر شیکاربی نے لی پا ڑب یکی طرف تی ربکا کا اور وہ کی شکارکو جا لگا تق امام ابو یسف تی E‏ 
میا ان شکارعطال ہوگاء ا ےت دش ھی سے مردی دوسری روات میں دو علا یں ہوگاءکیوکلہ ان 

یس فا تکل ے۔ 
اللََات: 

سک ھی طاجرادۃپنڈی۔ طذکاۃ 4ن ارق . 

اکر ال رف کی یڈ ی ہو اس کا : ۱ 

صورت لہ یہ ےک اکر انیس نے پ ا ٹڈ کی طرف تی ہیا اود یرک شارکو ات ا شیا ک تی صر اام 
ااوئیسٹف یڑ ے دوروا نیقی ںمنقول ہیں٠‏ ٭ 

(۱ دہ ارعلا ل سے کیک ھی اور یں سے پرا یک کار ے اناج طرع ایک گار رت کے سے دوسرے شا رکو 
لگ چا ےکی صصورت ٹیل دوسرا شکار علال ہوجاح ے: ای طرح صورت متت مل نج اور یکی طرف تراندازگی کے نے میس 
: دوسرے خا رکو تی رگن سے وو دوس را شکا ھی علال ہوگا_ ۱ 

(۴) دوس ری روات ہے س ےک نرکوارہ شکارعلا کیں موک > بوک کا رکی علت کے لیے ا کا مش رودا بالذ ما مون کی شرط سے 
اوبصورت مت یں بل اور ڑ ی مس زز شتوو ے اس لے شکارعلا ل کس مر »صاب E‏ 
ادر اوی تاق خان می ال ےی ون ےکی صراح یکی ے۔ ۵۱۰/0 ) 


کر گی ۔ ہی 


ولو أصَاب الْمَسْمُوعَ و ا ا لانه لامعتبر پر بطنه مغ تنه . 
تزچه: اور اکر تی رای کا رکوک ہین سکی 1ہ ٹ گن یی الاک ای نے ا سآ مہ فکوآ وی تھا الین ا تک وہ شکار لااو وہ 
علال سے وتگ شکار کے ن ہہونے کے بح دای ےگا نکا اتپا رک سکیا چان ےگا- 
ر 2 ا 

مورت مت ہے ےکہشکادی نے ای کآہ ٹک کن اے انا ن کہ ٹول یگ ربج ھی اس نے تر چلای اور دہ ت کی شکار 
کو چا لگا اور وو مگیا فو ا ورت میں شکارعلال اور ہا وگ یہاں ا ای کک یس تارٹش ے الا کا 
نل چوک صید بوا ہواے اس لال بی کا اتتبارکیا جا ےک اوخل کے اصطیادہون ےکی وج سے غکا رملا ل اورماح ہوگا_ 


و ا جلر(م) اھ لات نر EOE‏ احم غار کے جیان ٹل 6 


کا گے ىس 


7 6د »5 ور و ہو 
رادام عى شر و سی و سے بد وی سپ لت 
فتشترط السهِیَة عند رمع لن مَکَلٌ لھڈ الع يِن الاق رلاب مِنَ الْجَرْح لَِتَحَقَقَ مَعَْی 


الّكَاۃ على ما اه . 


لھا : اور جب قاری نے ت راٹدا زی کے وت تہ بڑھا تذ جس ظکارکوت رگ ےگا اس ےکھایا ہا ےکا بش رط تیرنے کیا ہو 
اور( ای ٹم E‏ ت ر کے ڈ ر یج و کر نے وال ہے اس ل ہک ترذن کا آ الہ ےہا گے کے ون 
مشٹردط ہوگاء اور شکا رکا ہن قنع کی اس ئل سے وزم گا ضروری ہے تاک زا تکام یق ہوجاے ا تفحبیل کے 
مطابی سےکم یا نکر ے ہیں۔ 
تیر چلاتے ونت یم الد پڑھنا: 

مورت ستل ہے ےکر ولوار اور ارا کلپ کے ذر یچ شک رر نے کے لیے رسال اود ھی کے وش نسیب ش رط سے٠‏ اب 
الرکو قش تی پا مجر سے اور وہ تی کی شکا رکون کک اسے کردا ہے اور اک نظ مکی وجہ سے شک ری مورت موی ےووہ 
خا رعلا ل اورمباح ہوگا ول ہرز کا آل ے.بذا تیر کے ذر لیے شک رکرنا وریت ترے فا او رر ےنکر 
کی سورت می شا رعلا ہے اذا تی مارکر ھا رک کی عصورت م بھی شک رعلا ل ہوگا واو وہ تی شکار کے بدن کے کی کی جے 
یس گے کیوککہ ذکات افطرارکی میس شکا رکا دا نل فنع رجتا ہےءلہنرا بدن کے جس ےی مک جاے کا زکا تتن 
0ص 4 


ے پر اس و لئے EEL‏ 


قال فان ادر گۀ حا دُكا٥ء‏ رقد تناها بو جُوههاء وَالخِْلَافٌ فَبْهَا في الفضل الوّل فاد ميد 


زچه: فرماتے ہی ںک چ راگ کا ری نے شکارکوزندہ پال افو وہ اسے ذ کہ سے اورم اس من اوا کی تلام سوراڑ ل میت میان 
کر که ہیں اوراس میں اختلا یکو یی ل میں یا نکر گے ہیں نا ا کا اعادو سک گے۔ 
ارز نول جاۓ لو با تقاعدہڈ ضروری ے: 

ورت ستل یہ ےک ہاگ رتیرانداز کے تی رسے شکا کشم کا کان اس زم سے ا کی مو ت کی ہوکیء بلنہددہزندہ گیا اور 
زتدہ شکادگی کے تھے لآ یتو اب اس شکار کی علت کے لیے اسے رن شرط سے اور برو فنع ال می عل تگال پا 
گی A‏ پرل ن ذکات اقطراربی کے زر یج قصو وکو ما لکرنے سے ممل اکل کن کات اغتیا ری راد ہدگیا ہے 
اس لے ضا گے کے مطابی اب ال ےن میس ذکات اقتیاری جن ے اور برو ن جانور علا لکیں ہوگاء صاحب تاب 
فرماتے ہی ںکہما نل یس پوری دضاحت کے سات م اے یا نکر کا لے ہیں اس لیے اس کے اناد ےکی چقدال ضرورت کیل ے۔ 


و و وی 


7 ىح١‏ حصح پر و ا ا ر $ 9 
راا وقح الهم بل فحَامَلَ حت عاب عَنهوَلمْ بر في يہ تی اَصَابة مء ال وان فع عَنْ 


شی جلر(م) PRIOR‏ ےکی یا اکا م ار کے میا نال ۶ 


لبه م أَصَابَه م مالم يوگل ماروي عَن٭ الي عَليه السام انه گرة اكل الصَيْدِ إا عاب عَنِ الرَاِي 
قال لعل هوام 1 فک ر عر ر رک فا ف کس یج ر رن 


ر چہ: نے ہہ سکہ جب تی کا رکو گا کین پھر مقت کے اتی د دائ کےا ہوا ہا ںک کک فکا ری سے اویل ہ وکیا اور کا ری 
برای راا کی تلاش یں گار ہا یہا ںک ککہاسے مردہ پا لیات شکارکھایا جا ےکا کی کر شا ری ا یکی جلاشش سے کیا ا 
و شکار لکھایا جا ےگا ال عد بی ٹکی وجے جآ پٹ ے تقول س ےکآ پا سے اس شکار کےکھان ےک وکرو کچھ گے جو 
00 ۴۰۰۷۷۷۷۳۳ 
دوسرےسبب سے مو یکا ال موجود ہے اذا متاس ب نیس ہ ےکہ ا لکاکھا نا علال ہو یرتک اس باب میس ار موہوم ام تق کی 
رح ہے اس دک لکی دجرے چو ہم روای تک کے 
اللاث: 

الپ اپآ پکوشقت او لف میں ڈال ے۔ واک را حشرا ارک ےکڑے یرد امم 
دہز کا یت کے شد اورا ہت شد و ہو 
@ اخرجہ ابن ابی شیبۃ فی مصنفہ فی کتاب الصید باب الرجل یرمی الصید و یغیب عند حدیث رقم: .۱۹٦۷۱‏ 
اگ رشکارنظروں سے اویل ہہو جا ےلو اس کا 

مورت متلہ ہے سب ہک ران داز نے شکار رج رچلایا اور وہ شا رکوزگا کی میان شکار برا ںکاکوئی ناس ا یں موااور شکار تر 
نے کے پجھھ للع اعد شقنت انل کےا وااو رخکار ی کی نتر وں سے اویل وکیا تو اب ال یکی دوصورتیں ہیں _ 

() کار کے ناب ہونے کے بل اگ غکاری نے میں پارکی اور وہ پرستور ا کی حلاش و ہجو بیس لگا ریا ء پال ی کہ 
9 ساد ا 
ل ےک شیا ریک مل ات ملا کنا اوراس کے علاو کی دوسرےکام می شغول ت ونا اس با کی علاصت س کے دہ شگکار ا کی ۱ 
ہوں کے سا سے بی مرا ہے اور ا کی موت اک کے تیرسے موی سے اس لیے ا ےکھانے می کو حرج یں سے۔ 

(۴) دوس کی شکل ہے کہ جب ششکارتیراندا زکینظروں ے ناب ہوا نو ووی تنک پا کر ہی گیا اود ال نے اس شکارکی 
رش وع لوی ینوی دکھائی لان بچلراچا تک وہ شکار اسے مردہ ہم دست ہوا ا کا حم ىہ ےکا ےکن ںکھاا ہا ےک 
کوک ہآ پ نف نے ا سے شک ر اھان اکرو چیا سے او رکرااہ کی قلت بیقر اردکی ےک شایدڑ ن کے چانوروں میں ےکی جاور 
نےا ےا ار در دا ے درا ےا نرکھانا ھی ہبتر ے۔ 


Ler ARL SDS ج ناب‎ 

ولآن احتمال الخ برصاتپ براییک o‏ نپ کن خود نی اکر کا کے فر ما کرای ےت وا وی 

شال ہے اس لیے اسے علاحدہ ا کہ ےکوی مان ضرور ت کی ی »کیو بس بآ رکا سب ےلوک ضرای هوام الارض 

یہ رمال صاح کاب نے بسب بآ فخرکوعل تم قر اردیا سے او راہ چ غل ت موہوم ہے مین سیر کے باب میں ووت کی طرح 
سے اا لی کل خانی میس شکا رکا کان ی اتر ے۔ 


٤و‏ و 


الا آنا اَسْقَطا اعبار ةمام في لبه صَرَوْرَة أن لایری الإصطياد عَنهء وَلَاضرَورَة فيم إا لع عَنْ لب 


دے ار رو 7 : 7 د 
لی ور یرن سې ټی الذي روَا حُجَة على مالك مويه في گول ان ما اراي 
او ب ہو 


نه اذ شا ئن تع قدا بات َة يحل . 
رچه: کن ج بتک شکارکی شکارکی ٹب بی ہوا وق کک ہم نے موہوم کے اتا رکوسا ق کرد ی ای ضرور کی وچس ےک 
شکارکرنا ای سے نای یں موتا کن جب شکاری حلاش سے بی جا ت کوک ضرورت نی ے >کیوکگ ای خویو بت سے انز از کان 
ہے جو شکارکی کے کی کےسبب ہوہ اور مارک روا تک دہ عد بیث امام ما کک واوا کے خلاف ان کے اس قول یل جت ےک جو غار 
شکاری سے پیا ےار دہ رات نگ ار ےا علالی ےکن اکم را گے ارے نے علا یں ے۔ 
اللغاث: 
یع ری 4 نال ٢ون‏ فار موا ۔ الح رز 4 چنا۔ لتوار یٰ4 ججنا۔ الم ببت که را تی ںگز اری۔ 

ایک اشکال اورا کا جراب: 

ال عپارت بی درتخیقت ایی سوال مقر رکا جواب دیا گیا ہے سوال ىہ کہ بقول آپ کے جب صید کے باب س 
امرموہوم ام شف کے در ے میں سے و 7 مور شی کے ما ا کرات اھ لے بھی سے 
علا ل ونا چاہے مکیوکہ ا ورت می بھی یو ہم با ہےکہاسے ہوام الارض ےکی موی اا وتم کے کیش نظ راس 
صورت می ںچھی علا ل کں ہو نا چا ہے الاک ہآپ اس صورت میں اے علال سک ہی ںآ خر ایا کیوں ے؟ 

صاح کاب ا یکا جواب د ےت ہوتے فرماتے ہی ںکہ بھا یا ہرکا مکی گند گے عاجت اورضرورت رہق ے اور ”الضرورات 
تبیح المحظورات“ کا ضابط آپ بہت لہ سے پڑت کے ہیں ءلہذراائس صصورت شی اک ضرورت قت م نے مہ صل 
کیا کہ ج بتک غا ری خا ری طلب ٹیل ر ےگا اس وق تکک کم مو ہوم کے اعتبارکوسا اش ارد ہی کے یوک کار مو ا ایا 
موتا کہ جانو زم کے کے بح کی مھا ڑ کی و یرہ یی لوگ اا ہے ادر ا سے کل کر نے میں وت ت گلا ےہ اب اگ ہم تکار یکی طلب 
کے پاوجودشکارکی اوی کی تیو یت پر اس کے کرام ہو ےکا فو کی اگادمیں کے نذ پچ راصطم رکاورواز دی بتر ہو ہا ےگا اور کار یکی 
سارک تحت پہ پا فی ھر جا ۓگاء ای لیے جب تک فا ری شکا رک یہو یش ر ےکا اس وش ت تک ام رمو مو مکو اق ھا جا ۓ گا ال 
جب دہ خا رکا ھا چو د ےگا و چرام مہو مح رہوگ ءکی نہ انس صورت کل ا سے سا ق اکر ن ےک یکوکی ضر ور تکل ہے؛ ای لیے 


لو نابا بلر) پل بی SEBEL‏ ا ہام شاک انام ا 
کطلب سے رکنا اب غکاری کے ال اور سے ماک ےلپ اس ےم خی ررد ےک یں چنداں رور یں ہے 

والذی الخ ا کا ماگل ہے س ک راما م ما کک وای فرماتے ہی یکر اکر کا رک سے ناب ہے کے بحر کارا کی اک 
چگ زار د ے اور یمر لے و علا ل یں ےکن ار دہ راگ ارنے سے پیل یئل ہا ے تو علال ہے ین اھوں نے صلی 
وقرمت کے مال رام گن ار نے اور گار ےوعد فاصل تر ار دیا سے گرا نک فصل درست ہے وگ ما رک میا نگردہ 
مث یں ملق ”اذا غاب عن الرامی“ ے اوراسل یل رات دخ رہگ ار ےک یکو تی یا شال ے۔ 


sss, ت‎ 


وو وج به جَراحَة وی جَرَاحَة سهم دحل له ورم مکی الإ وراز نه اتر مُحرماہ لاف 
وهم الهََام» وَالْحَوَابٌ في رسال الگلب فيٰ هدا كَالْکوّاب في الرَمي في جَمِیْم ماد گر ته. 
تنجد: اور اکر تکار نے اپنے تیر کے نشم کے علا وو شکار سکوی دورازقم پیا تو وو عطا لنیں سے کیوکمہ بر ایا و( ےن 
سے رازان ےہا ا گرم شارکیا جات ےگاء برغلاف موام کے اور اس سللے میں اسا لکل ب کاو یحم ہے را یکا ے ان 
تما صسودرقوں میں ٹیل چم نے جیا نکیاے۔ 
اللغاث: ) 
ط(جراحة زلم سهم ) تر هوام )راث الائشل۔ فآرمی 4 تراندازی۔ 
حب شکار شی مورت کے دوس رے سب بک اشال ونو صلا لک ہوگا: 

سورت ستل ہے ےک مان میں بیا نکردوتخصیات اس جال سے تخا ق یں جب شکار س قاری کے جی رکے علد ہو 
دو ازم نہ ہو کن اکر شکار یں شکارکی کے تیر کے علادد دوس بھی زم مونو ای یل فارطا لال سواہ دوسرے نت مکی ہونا ایک 
ایا وم ہے جس سے کا رکا خالی ہنا کن ے» اس لی ےک پمیشہ اس مس ووسر میں کنا اڈ اس وہ مک اتا ہوگا اور چوگگ ہے 
معا مل رم تکا ےا لیے جانب حم تکوز ا ہوک اورشکارترام ہوگا۔ 

اس کے برخلاف وام الاش کے وہ مکا لہ ہاو وہ اس سے اح ارک نیس ہے اورشکا رکا ز لن گنا او چوا مالا 
کا سے نگ کرد ینا مو ہوم ہے اس لیے یہاں شکار کی طلب اورعدمطلب کے مطابق فیصلہ ہوگا۔ ۱ 

والجواب الخ فرماتے ہی ںکہ مرکودہ تلا م سورت ں میس جوم ری اور تیراندازئ یکا ے ویم ارسا یکل بکا بھی ہے یجن 
شکا رکی طلب اور عدمطلب کے موا نے سے ر کی جن جن عورتوں بی حلت او ررم کا عم ہے ارسا لکل بک یبھی اک صورتڑں 
یں عات وترم تکام گ ےگا 


ہے ےر ب ل مر وھ سےے . کر ور ےہر رم رد ٤ور‏ لرل تو۔ کو ووو د 


1 ے3 ,۰ و کو ےس ے ا ٤‏ ر 0 ت تو >۔ کی کیپ 
َال وَاذَا رمى صيدا قوقع في الْمَاءِ اؤ وقع على سَطح آو جَبَلٍ ثم ترڈی ينه لی الارَضٍ لم یو کل ءلائه 
رس را رھ رر کی راو وسر ٹر روہ سو ا د ووو 8ا ہے كو و 3 
المتردية وهو خرام بالنص» ولانه احتمّل المَوت بغیر الرمي» اذ المَاء مهلك» و کذا السقوط من عَلوء 
ا َ‫ م سے کو وا 24 و 


9 الا جرم) ELLOS‏ اکم غار ے باعل : 


یوید 7 ¢ 0 س5 


بد ذلك قله عَليه السّلام ملعي ا وان وفع رمك في الما گا قا تال قانك لاتذري ا ا 


رہ روو 


لَه او سَھْمَكَ. 
چ4 : نر ماتے ہی کہ جب کک رکو ترادا اور تکار پا می لگ گیا یا چت یا پہاڑ ہرگ ڑا پچمروہاں سےلڑحھ کر زین کرات 
ا ےکی لکھایا جات گا کیوئکہ ددمتردیہ سے ہجویس ق آل ےرام ہے اوراس یک کرو تی رکے !خر مو تکا اتال رکا سے یوک 
ای یا پلا کر نے دالا ے اور بلندی سگرن بھی کک ےآ پ ٹف کا دو خر ان کی ا کی تا خی رکرنا ے جوآپ نے خضرت 
ع رک سے ارشھادفر ایا تیک اکر ہا را تیر ارا موا تکار پا فی کر جا فو اس نرکھانا یرتم یی چا کہ بای نے اسے ماراسے یا 
ہار ے یر اسے ماراے۔ 
اللاث: 
جراخ تم سم ےر لزا بنا۔ لرام رات ااش۔ ری 4 لزعل گرم ۔ 

السقرط بر عل بلندی۔ رم تی لگا جانور۔ 
تیج : 
ا 0 اخرجہ مسلم فی کتاب الصید, حدیث رقم: ۷۔ 
شکار کے تیر کے کے بحر اف ویره کر ےکا ٠‏ 

صو رت ستل ےس ےکا کی خکاری نے شکاد تیر چلای ادرت رگن کے بعد شکار پان مک کیا با کی چت اور پھاڈ وغیبردیر 
اکر ابچ روہاں سے مم ککر زین کہا مرا وھا نو ا کا م ہے س کراس ےکھانا علا لکد سے ؛کبونکہ می شکارمتردیہ سے اور ترد ہے 
ھی ں اق ٢ن‏ ےا م ادنجا ہے ہق رآ نکرمم نے ”والموقوذة والمتر دی والنطیحة“ کے قت ا یک رم تکوآ شیا راکیا ے۔ 

اس کے رام ہو ےکی دوسرکی وسک ہے س ےکا کی موت بی تیر کے علادہ پا سے ڈو بے او چت و یرہ سےگمر ےکا 
بھی پات رکا سے اور چوک ان اسبا بخان رمت سے ےہ اس لیے اھ یکو تر ج ھال ہی ء ا کی تا یآ پٹ کے اس 
فرما کرای ےبھی مون ے جا آ نے خضرت مرک سے ارشاوفر ا اک ہاگ رت پارا تیر ماراہواخگار فی کر جائے تو اے 
نرکھاناءکی ولک ہیں یہ یں ہ ہک د وق ہارے تیر سے مرا ہے با ای سے اورعدم اک کی توعلت 0 سے وی 0 
بھی ہےاس لیے جوم پان کا ہوگا وی مھت دوخی رہ ےکر ےک کی ہوگا۔ 
وان وفع عَلی رض ياء اگل نه لاکن لحرا عه رفي ِعیتَارہ سد سذ باب باب الاصْطِياكٍ بتعلافِ 
ماقم لله ن کن احور عَنهء فَصَارٌ الَصْل مت لْحَرَمَة رت اد ا وگن خر عَمَا هو 


ہ ود و رلور 


مبب الْحرَمَة تَرَجُم جهَة الحرم إِحَتیاطاء وان گان مما لَايْمن التحرز عن رای وُجْودة مُجری غذمہ, 


و ایل بل 0 صطر BERI‏ اکم غار کے پان یں 4 


دوو 


لان دن الَكلیْفَ بحسب الو لوسع. 
تنجد: اوراگ رش روغ ی می ششکارز مین برک گیا تو اس ےکھایا ہا ےک ءکیونکہ اس سے ہین من یں ہے اور پچ ےکا ابا کر نے میس 
کا رکا درواز وہن دگرنا ہےء برقلا ف کہ ی ورت کے کیو ای سے ایا یکن ہے اللہ می مکی کہ جب ملت وقرمت دونوں کے 
بب تع وچا یں اورسیپ رمت سے بین کن ہوا اعقیاطلا جااب حم تکوزر ج دی جا ۓےگی یکن اگ اییا سبب ہو یں سے بنا 
نا اک وہورعر “بب کے در ہجے میں ہہوگاء اس لی ےک نیف بز رسعت ی موی سے 
اللغاث: 

ید اء رون ےی سد ب ہک کا الاص لیا چو غا رک مصدر باب افتعال فالخ رز بچنا۔ 
فار کے فو رآ ز م۲ن کر ہا کا ٣‏ 

صورت متلہ ہے س ےک ہاگ شکارکی نے شا رکو بارااور وہ شکارز مین کر اور گی تو ہا ت اورعلال ہے ءکیوکہ شکا رکا ز لن ر٠‏ 
الیک ای یز ہے جس سے پنا ن ہےہ اس لہ نٹ مکھانے کے بع رکو شکارز ین ی کرت ہے اذ اگ م زین گے 
سے شکارکزترام قار یں کےا بر شکا رکا ورواز ھی بندکرنا لامآ ےگا جج بکہبعلال اودصباح کام اود ای یں اس طرحع 
گی پامندریاں عائرکرنا مناسبیں ے۔ 

ال کے برغلا ف اکر کا رت اور پہاڑ وغ رہ ےرتا ےا کہ معام ل شا وناور ہوتا ے او ت کا رنآ ہے اس لیے 
ال ے ینا نا کن ہوگا اور اس سورت یں عل کا شھوتئیں ہوگا۔ 

فصار الخ 7:7 ور لے ا و کے وھ ون 
کے سب مع ہو جا میں اورسب ب رمت ان چیزوں یش سے موی سے ا قاط دات ازنکن موتو اس وقت اعقیاط] پاپ حرم تکوت ج 
وی ال ہے تام اکر سیپ رمت ان ون ات وشن سے عازن زہ ہو اس صورت میں سیپ مت کے وچورکو 
اعدم شا رک ی گے اوراسل کے پامتقائل چوک عل یکا سیب مو جود ے اس لی عل کا فیصلہ صا درکرد میں کے ؛کیوئ اکر سیپ رعمت 
ےار Ey‏ کے پا وجو ررم تکا فصل کیا ہا ےا تو مکلفین کے سات رتح ری اور زاوی ن وی ملا کرم نے 
صاف نول مل بے اعلا ن/دیاے ”لایکلف الله نفسا ال وسعھا“ ت 


َه بیس رر سط رقع لی ارس ار راء رو لی جنل 
فترڈی من مَوضع الى رج حُتی ری ی رض او قوقع عَلی رمج مَنَصوْب َو قصَوٍ َة E‏ 
على حرف اجرولاختمال أ حَ هذ تله 

: تنم : برو بب نس ےا ر mT‏ کی ینف کر ارز یکن کرای کا رک نے اسے تر 
ارااوردہ (شگار کی پھاڑپرتھااوروالں سے لح ککر دوسرئی ز می نکی طرف ا مم کگیا یہا لک ککہ زین ہرگ کیا یا شکاری نے فار 


3 اک ابا رم ARM SES‏ امام شا ر کے مان شی جا 
کونیزہمارااوردوگاڑے ہے نیزے پہکگرا یاکنڑزے پانس کرای اہیتٹ سے ےکنا ے گرا یوک ہے ا تال س کان چزو لک دھاز 
نے اے مارڈالا ہو-۔ 
اک ار 
اللغات: 

مز .8 کر 7 ٠‏ وو 

سجر 4 درشت۔ الط ب4 دیا رکاوٹ۔ اجر بی ات وره طقصبہ پچ سرکنڈاء انس ارمح نجزا۔ 
ال ضا ی ےکی مز : 

ال عبادت میس ان اسبا بک بیان ہے جن سے ات اشن ے اور ان اسباب سے ات ازن ہوک دجہ ہہ ہ ےک عام 
طور پر شکاردرشت یا د لوار وره یس ما بلک کار ایا ہو ےش شکار نے شکار پر وارکیااوردہ شکارسی ررضت ارات 
گیا یاک ولوار یا کی اینٹ ےکی گیا ای کے بع دز ن کہا ا غگاد پپاڑ ے یٹ ہواتھا اور کا ری نے اسے تر مارا روود ال سے 
لک رزوی کا فان کے تزع بلک رایاشکاری نے نجزے سے شکار پر دارکیااوردہ شکار یکڑے ہو ے پڑے کرای 
کی بلس کرای انت س ےکنا کرات ان تام صورتڑں میس کا رن کھایا جا ےگا اور پاپ حرم کوت تی د نے ہوئے اسے 
ام ق رار دی گے ؛کیونکہ ان صورتڑں یس ہے اال س ےک شکار شکاری کے وار سے مرا ہو اوران چیززوں یش سے کی وسار سے 
ای موت ول ہے اس یی اس اال کے ہوتے ہو فا رک عل یک فم سکیا ہا ےگا۔ 
وما لذیمکن الاحتراز عَنه اذا رقع على الذرض کما د رتاه او على ماهو فی معنا كُجَمَلٍ او ظھُر بي 
گے ےو 2 دےے لے ڈرو ے و بر وہ ےج ی عق رص گ5 ہ۔۔ 08 
او لین موضوعَة او ضخرة قاستفر عليهاء لان وقوع عَليه وعلى الارض سواء. 
نیا : اوران اسباب میں جن سے بھا وخ یں ے جب شکارز کن کے لیس اکم نے میا نکیا ی انی چ کہا جوز جن 
کے میں ہو کے پہاڑگھ رٹ چت با یڑک موی بی اہین باچٹان اوردو شکار( یں پرگرا)اسی پک گیا ہکیونہ کا رکا اس پراور 
زین کر نادولوں برام ہیں۔ 
اللغاث: 
طاجبل ہ پبان۔ طهر )تهت ۔ ابنة) امت وإصخرة )چان 


تونح: 

ال عہارت میس ان اسبا بکو با نکیا گیا ہے جن سے ات از اور با وص نیل ہے کے پپہاڑ ہر تا راکنیا چت با نان 
نرہ کن اور برو ہیں تم ہوچانا ت چوک عام طور پر شکا رآ چیزوں پگ رتا سے اس لیے ان سے ات اکن یں ے اور ای عدم 
اڑا زک بنا بر ان صورتڑں می فک رک عل یکا فیص نکیا گیا ے؛کیوکلہ پہاڑ اود چنان بر شکارکاگر نا ورز ن گرا دوفو برای میں اور 
زین پرگراہواشکارعلالل ہلیذر پھاڑ وی رہ گرا ہوا شک ری علال ہوگا- 


SOS O Hl‏ ےر OER‏ ہار ماش ےم 


7 ا TE‏ و EAT OT‏ 2ص 2 سے س۶ ےر ا 
وذ کر في المنتقی لو وقع على صخرق فائشق بطنه لم یوکل لاحتمَالِ المّوتِ بسب آخرء وصححة 
۳ سم وام َ‫ ص ص سے سے 
الخاكم الشھیدء وحمل مطلق المَرّوي فی الاصْل عَلى عير حَالَة الانِقاقء وَحَمَلَه سمس الم 

7 4 ڈذے راا ا ا ور سر 
السرخيي ايء على ما اَصَابَةُ خد الصخرة قان بَطنه بذلك وحمل المَرُويٍ في الَصُل عَلی اه ل 


يه من ال رة[ مايصِيبة من اض لو رقع عَلبهاء وذلك عفر وها اصح . 
تزنچمنة رش ل ہے بکد س ک اگرشکار پھر ےکا اورا یکا پیٹ بی گیا ا ےک سکھایا جات ےگا ءہکیونکہ دوسرےسبب سے 
مو تکا ال مو جود ہے اور حم شیر ولچ نے اے جع قرارد یا ے اورم سو دکی ملق روا کو پیٹ کے نہ پیٹ ےکی عالت کو ل کی 
ہے اورٹس الام نی ای نے اسے اس صورت رو لکیا ے سے برک ا دج سے شکارکا پیٹ بین ٹ گیا +واور 
اسو کی ردای تکواس عاللت رمو لکیا ہ ےک گی ینت سے شکارکواتی ی چو ٹکپٹی موی اسے زین ےکپچ اکر دہ زین بر 
گرتاء اور مقار محاف ہے اور ےا ے۔ 
لچ اڈ کہ کپ پت ہیں :اھت ۔ وة 4 ات ۔ صخر ان چھر اسيا رکھب جانا۔ 
پچھ رگ ےکی سورت سس فصل : 
صاح پ کاب نے ال عارت می حاکم شی اورعلا مہم شید و کے ےکن اتو ا لک ہیا نکیا ےکا عاصل یی ےکہ 
اکر زم گنے کے بعد شکارسی بتر برگرا اود ا کا پیٹ چ گیا ت ا یکا اکھانا علا کیل ہوگا کیرک پیٹ کم کیا وج ہے اس کار کے 
دوسرےسبب سے مرن ےکا اکال ہوجو سے بی ما اکم یکا ٹول ے اورعا ا ہے اس تو لوی شراردیا سے اورال کے پالتقائل 
سوہ میں چومضکق یہ گیا ےک اکر بر بر شکا کرات دہ عطال ہے ا قو لکو مام شی نے ا سورت کو لکیاے جب ر ر 
۱ کر کے بعد شکا رکا پیٹ تہ کٹا ہاور ظا پر ےک جب ا ںکا ".و کے تو رور ےسب سے ای بے مرن کا اتال مخ 
ہوجا ےگا اور شکار ی کے وار سے ال کا مرا کن ہو جات گا اس لیے شک رعلال ہگا۔ 
سمل یک طرف ےل جے: 
ماشہ کے بالنقالی شس الام می نے عاکم شی کے اس فرما کرای لووقع على صخرة فانشق بطن وای 
سورت بو ل کیا ے جب شکا ہاو رکی وصا ری ہواورای کے نیج نیس پیٹ پٹا مو اورا یکی موت وا موی ہہ مھا ہر ےک ای 
صورت می کار کے زم کے علادہ دوسرے سبب سے مور کا اال یں بللہ شی کی سے اس لے اس صورت میں نے شکار 
کا تام دنا نگ ہرد اہر ہےء اس کے برضلا فسوی میں امام ویڈھیڈ نے جویملق عل تکام ایا سے دہ اس عالت مول سے جب 
ابینٹ اور پر ویره سے مانو وای بی چو ٹف یی موی زین 090 سن اور نلاب ر ےک ز مین سے کے وای 
چوٹ معاف ےلپ زا اگ اک منقدار جس چو ٹ کی ہے ووی سحاف موی اوراس چو ٹکا شکارکی علت ےکوی اش نیس ہوگا صاحب 


ج SARL DIRO HU‏ عسس 
دای اه ا ی چ صدا ہے ہکیوکہ ای می کے اور نہ کے کے درمیا نکی فرق اورتا وی لکی ضرور یں ہے اور 
صا ف سیر ھا سل ے۔ 


زان گان الک م کن گات اجرح یسل فی اء اکل ران عست لا گر كارا زع في الاو 
رجه ادگ فدہ لی ہو کرشم پالم نہ ڈد ی ارکھاا ہے٤‏ اورک یم پا س ڈو ب ہاسے کی ں کیا جا ےکا 
جی اکا ی صورت میس جب شکار پان لگ گیا ہو 
اللغاث: 

ای چہ نی میں رنے وال ی الجر اخم انعمس ناء ول ناء ڈوبتا۔ 
صو ر ری مسیلے: 

فرماتے ہی ںک شیاری نے جس شکار کیا ےاگر وہ شکارکوئ یآ لی برندہ ہواورزم گنے کے بع را کا زم پان یش ڈو یا نہ ہو 
و ا ےکھایا جا ےگا یوک اس مورت ٹیل ال کے زم سے مرن کالیقین موگااور پاٹی یرہ سے ا کی مو کا اع م ہو چائۓے 
گا ہاں اکر شک رکا زم ل یں ڈو بگیا تذ اب ا ےئ لکھایا جات ےگا کیوکلہاب ہیا تال دا ہوگ اک ہا لک موت پال ٹس ڈو بے 
گی وجہے مو ے اور اال کے وت ہو ۓے حا ت کا ٹیم سکیا جا لت جیا کالہ جافور پال می کرک مرج ہے دو علالئیں 
ہو اک طرح صو رر مست کی شک چان می ںبھی انو رعلا یں وکا _ 


ا ا اا ےک کا کرد کک ا ل کل الک ف ات که 
ال ساب الوعراض بعرو آم یوگلء وان جرح یو گل قول عليه السام فيو (رمَااصَابَ يحَذّم 


چرھہا ا 


َكَل رم صاب بعَرضه قلا تا کل)) وله ابد من الجر ح لفق عى الاق على مَاقَدَمَاه. 
تنجد: اور وہ شکار جصے اتی ڈ ت ڑی کے اتی ای پل والا تی لگا ا سے سکھایا جا ۓ گا اور گرا سے زیکر دیا کھایا جا ےگا ای 
لی ےک محراضش کے سال می سآ پ کا کا ارشادگ را بی ےک ننس کرک دھار کے س ات تی لگا ا ےکھت اور تے اپٹی ڈ نی کے سات کا 
اسےم کیا اورا س ےک زی رتاش رط سے اک کات کے مت یتقق ہو نہیں ءا تخل کے معا بن مس ہم پیل با نکر کے ہیں ۔ 
اللات: 

معراض ہ ےک لک تیر پاعر ض 4 ڑا کی مت ۔ 
تضنح: 

صورت متلہ ہے س ےکر وہ شکار جے اخ ریکل والا تی لگا ہو اور ای تی رکا سا حے والا حص یں گا کک ورا کے ےا ے 
تی سکھایا جات ۓےگاءکیونک علب صید کے لیے ذیات شرط ہے اور کا ک قن کیل رار تیر سے موک ی خی پل والے تی ر کے سا نے 
سے کے سے ہوک اورصورت ستل یس چوک ہت کا درمیالی حصا ہے اس لے اس سےا نا چھوڑن تق ہوا مین زک تق ق نہیں 


کم وی ال 


9 و ایا IYER‏ سوج رےعععیدصض 
واوو چ 6 موک پھر شیا کی علا یں ہوگاء ای لے عبارت کے اگل ججز ء یں نر مایا کار تیر شک رکو زی 
کرد ےا شکارکھاا جا ۓےگا کیل ال صورت می ذکا کا کی شی ہوجاۓےگاء اور بھرتضرت مدکی بن حم اد کی حعدی کا 
مون ماأصاب بحدہ فکل وماأصاب بعرضہ فلاتا کل ( سن جس شک رکو تی رکی دھار گے اس ےکا اور کے ا یکی ڈیڈ ی 
گے اسے م تکھا بھی نی شد کر ک ےکھان ےکی عت یکو با نکر ا ہے بس سے اس من اواو یھ یق تل ر* ہے۔ 


ال وگل مَاَصَابه الْندقة َا بهَا ھا تد َير وَلَانجْرَحُ فَصَارَ کَالْممْرَاض إا لم َخرقء 


کے تم ا ا کا ارا اق لیڈ زه نا ونیک قله فدہ 
ر گان الک ع ری ج بل کی لزت بجی > وان الْحَجَر حفيقا وَجَعَلَه طریلا 


E 0‏ 4 و ر وو 


1 وبه دة فَإنه یل > لانه یقتله بجر حه . 


تنجچے: فرماتے ہک وہ غار لکھایا جا ےکا صے غل لگا اورای وچ ہے ا لک موت موی کیونکہ ف ونا ہے اور ڑتا ہے اور 
زیسک رج اہن وہ خی ریکل وانے ت کی طرخ ہوگیا جب دہ اثر ہگھے اور ا لیے بی اکر پچ رین ککر کار ارا اور ای ہی اگ پھر 
نے اسے زیکر دیا فقا کرام نے فر ایا ہے ا یک ادل بی ہ ےک جب دہ بار مداو رای جس دھار ہوا اعا لک وج ے 
کر نے اپے بھارگاپ نکیا وچ سے اھ لکردیاہو۔ 

یٰ۳ "۹۹+۰ 0" ہے او گر پھر اکا وکن تی 
طرح اسےاسباہنارکھا ہواوراس میس دصار موز شکارعلالیٰ ہے »ہوک ےچ شک روا ہے زم سے ماردےگا۔ 
اللغاث: 

لیئر شب ایر ل کا تر عرض 4 چڈ اء چوڑا حص خد 4 دھار۔ البندقه چ فل مل ود4 
دبا ناءکڑٹا۔ اج تیزی۔ 
0 سھاز گاپ ا 
بندوقی اویل وغیرہ سے شا رکا : 

مورت ستل یہ ےکی شکا رکیل اورقا ای بترو یکا پھز و اورا سک یکول یکی اور ای ت یس شک رکی موت موی تو 
ا ےگا علا یں سے کیہ شیا رکی علت کے لے یکر شرط ہے اورف وغیرہ شگا رکون ڑتے پھوڑتے و یں کان زی یں 
کرتے :اس لیے ریکل والے تی رسے ایارک رن ےکی ط ررح وکیا ادراغی بل وانے ت کا شکارعلالینیس ہے اذا را رھ رہ سے 
اراہواشنکارنگی علا ل یں موا ٠‏ 


7 اکا جلر(م) کے ہے LOL‏ اجام غار کے ان مل ۹ 

وکذلك الخ فرماتے ہی ںک۔اگ ری نے پچھ ھی کر فار مارایاکسی پھر سے کک رکش یکی تو دونوں صو رتڑں می شکا رحلال 
سن کل کر کس رت ا اکر چ راک یل دصار م وکوت پھر 
بھی پر کے بھا ری ان سے ا کے مرن کا نال ہے ادنا چ کہ جب دوسرے جب سے مو تکا ا شال مو جود ا را سکو 
طا لس قر اردیا جا ٣ا‏ ۱ 

اس کے برغلا ف اکر بر ہکا ہواوراسل میس وحار ہو شک رعلا ل ہوک ہکیوک اس صورت ٹیل دوسرےسبب سے مور کا اتال 
تفع ہے اورزشم سے اکا مرنامصتنین ہےء ای لیے دہ علال ےکی ط رح اکر پھر پلک ہوادر تی رکی ط ررح اس ےلاک ررکھا ہو اور ای 
یس وار مونو بھی علال اورم باج ہوگا ءہکیوکنہ اس عصورت می کی ہے بات سن س کہ دہ شکار جاور کے تم سے بھی مرا سے اور 
دوسرےسبب سے ا کی مو کا اشمال گل ے۔ ْ 


وو رما برو حيو وَلم بصع بضغ ليجل ل قله دہ رگد إا َم با اب یت 


رو دے ےپ شا ےل ےل ر ا ات ت قل ق 
أَوَدَاجَةء لان الروْقَ فطع بعل الْحَجر گما تنقع بال فوقع الشك ار 


تنجد: اور اگ شکار ی نے شکارکودحار دار سیگ مردہ یھن کر بارا اور ال کت ئگ ای 
نے شک رکون کر مارا ے اورا ہے بی جب کا رس مرو کےا راو کا مرھد اروا ا کی رک کات سی کو کی پر 
کے ھا نکی دج ےگ یکٹ بال جیما کک سے ےم ںا( موت یپ شک دا وکا شا یں کے کے سے پیل 
بی شکارم کیا ہو۔ 
اللَغَات: 

مر رة تک مر وه دعارک دار ٹالم تبصع ےک ےا لکیا ۔ لان پچ جد اکر دی کا ٹک رید وکر 
دیا۔ اعروق رسالاو دا ج رک جو کے اورکرون یس ہوتی پش رگ ویره ۔ 
مار مز سے شرکا رکا 

ورت ستل یہ ےک ار کی ی نے مروہ نای دسا داراو رت پچ بین کر شکا رکو بارالن اس پھر ہے کار کے دن 
جس ہیں زغ نیس لگا اور شکارم گیا تق وہ علا ینیل ہوگا کیرک شکارکی عات کے لیے یکرت شرط ہے اور یہاں دوش رط عدوم ےء 
کوک فگار زغم ے کی٠‏ با نے بپھاڑنے سے مراے اک طر غ اگ ری نے پھر ھا ورس سے ششکارکی رگی ںک یں نو بھی 
کا رعلا لکیل ہوگا تاا لک موت یس شیک ہے ادراق طور سے یی معلوم ےک شکارکی کی پر کے نشم س ےکی ہیں ما اس 
کے بھارگی پیت سے اس لی ےک جن طر کا سے سے رگ کی ہیں ای رع پھر کے پھاری بن ےک کٹ انی ہیں اپ تکار یکی 
مو کا سب ب ٹین ئیس ہے اس لیے ا یکی عل ت کا فیص لک کیا جا ےگا۔ 


ل e‏ "مسب 0 و 


ور ره بَا ربعو حتی قله اَل 7 


ئل ان اله 
ےپ م ا و کو ابی کر رگن 2 
مات بالج . او بالفقل گان حَرَاما ِحَتَیَاطا. 
تر چه: وو راک کا رکو زی اککڑی ماری یہا ںک کک مار ڈ الات کا رحلا ل یں ہوک ءکیونہ لای شکارکو بوچھ سے مار ےہک ی 
کر کے کر جب اس یل دھارہواوردو غار کے یرن کات د ےا ان وش (از ےکھازنے شی سن کوک ضز یں سے کو (اب وہ 
ای )واراور یزے کے ور ے میں وب 

ي۶ى و" 
کی طرف وب موی نو شکارترام ہوک او راگ( موت کے علق ) شیک ہو ہے ادد :معلوم ہو کک شکارم سے مرا ہے یا ہو چھ 
سے تو کی احقیاطا رام ہوگا۔ 

عضا لیڈ ا لعز د پولھڑی- ا السیف وا شر ال مح چ یزہ۔ 
اک وغرہ سے فا رک ) 

صورت ستل یہ ےک اکرش نے اشیء ٹڈ ظا او تچ ربی وخر ھی کک غا رکو بارا اور خا رع مگیا تو ا ےکھان علا ل یں 
ہگاءکوئہ لای وغیرہ س ےمم جوموت مون ہے وہ ال کے بو چھ اور بھائی ی نکی دج سے ہو ہے اور ش یکر نا نیس پیا چاتا جب 
ک شکارکی صل کے لیے ا سے زکرم رط اورضروری ےہ ہاں اگ ری لای ےکنارے برک ویر و کی ہو یا اس میں جرت اور 
وار ہواو رپچ راس سے شکارکو مارک رایا جائے و اب وہ شکارعلال اورمپا ‏ ہوک ءکیونکہ اب اس انی سے شکار بارت اور تی گار ے 
بارت وولوں ام ہیں ارتام سک تیر وگو ار اورنیھزے سے مارا ہوا شا رعلال ہوتا ے پا نی رن ار کا رسای 
اور چا ہوگا_ 
ان سان میں اگل ام ضابا: 

والأصل الخ صاب باقر مات بک ای رع کے مسسائل میں حلت وقرم تکا یس لے کے ب ے ہتراور 
آسان فارمول ہاور شاپ ہے ےکی طور ر ھا رک موت ڑم سے ٢و‏ ے ددعلا ل ے اور جو قاری طور شل اور بے سے 
مر ہے دہ ام ہے اور سکی مورت کے تا یجنک کہ ددم سے مرا سے با بوچھ سے د کی رام ہے یوت فق ہکا ہے ضا پاد بہت 
مبور ہے "اذا اجعمع الحلال والحرام غلب الحرام“ ن جب کی ستل میں علا ل اورترامکااجشا ہوجاے برام ی 
کور یع ہو ہے۔ 


و ا جلر(م) بے ہے اکا م غار ہے ماش ۹ 


ہی ا و ا سپ کے 1> و پا ند ٢‏ 
...وی ڏه فَجَرَحَُ حَل, وا AE‏ صَابه بَا الي ار شض السَیْفِ لاحل 


گے ےسوں وو ے موی رد ر 


لاه قعل دَگاء وَالْحَدِیْد وَغَیْر فيه سَوَا2. 
تنجدە: اوراکر شکار لوار یا ری می اور ووک رکوا نی دصار ی طرف 5 0 مال ہے او اکر شک رکچ ری 
کی بش تک طرف ےکی با نلوا رک لکا و کا رلا لس ہہوگا یوت ای نے ششکارکوکو کر ماراے اورلوپا یرہ اش نل براجہ ہیں۔ 
سیف وار [سگین € ری قفا ) پشت ای جانب۔ و[ مقبض 4 دستہ ت طدق 4اونا۔ 
تچمری ب لوار ین کک ر شکا رک رنا: 

ور مستلہ ےک اکر 7 می سے وار ا ری کی کک شا رکو بارا اور وو شکا رکو گیا اتی رو وار لوار وسار 
طرف ےکی فک ال نا yy‏ ے کوک پشت 
انتک طرف سےگنا ای با تکی وکل ہ ےک شگاد بوچ اود پھاری ہی کی دج سے مرا ہے ادزم س ےنیل مرا ہے او اہر ہ ےک 
عحلت صید کے لیے زم سے ا کا مرنا ضر ورک ہے۔ 

والحدید الخ ا کا اکل یہ ہے کیل ار اور بالدق میں عحلت وقرمت کے جوالے سے لو پا اور یلو پا ولول پرابر 
ہیں میتی اک رلو سے ےغار کیا ارش سے وہ مرتا ےو کا رعطال تج ےو عطال ہیں لت 
ول رمَا فجَرَحَة وَمَاتَ بِالْجُرُحء اِنْ گان الجرح مَدمی ي ر بالإتقاقء وَاِنْ لم يَكُنْ مُذميا قَگذلك عند 
عض الْمَأَحَرِینَ سَوَاء گات الَْرَاحَة صَفْرَة او كير لن الام قد تبس بيت الْمنقَةٍ أو غِلّظ الام 
وَعند بعضهم بشترط الذْمَاء ق عَليه السلام ((مَاانھَر الام وَافری وداج فگل)) شَرَط نار 


سے گا ےد 


رجن بهم ن گائٹ کیره حل دزن اوتاه ون گا مَدْرَا بب لذت ولزذتج ا ولم 
تيل نه اله فيل اتل وفيل تل َء وجه القَولين دَعَل فما كرتا وَاِدا أصَاب السَهْم طِلْفَ الصيدِ 


زم عو کے سب یں لور رد۔ ہے وم و 


و قَرَنَه قان أَدمَاهُ حل وال لاء رھدا يوید بعص م 
لی : او راک شکارکو تی مارااو رت نے اسے زیکر دادرز مکی دج سے شکارم مکی تو اگ رش خو آلو ہوا بال تاق شا رعطال ہے 
اوراگر ڑم خو ٦‏ لوو ن ہوتو تش متا بین کے یہاں بی کم ہے واو نم بڑا ہو یا پچوٹاءاں ہک سوراغ کے گنک ہونے یا خن کے 
گاڑھا ہون ےکی وچ سے خو بھی رک اتا ہے اور حفرات کے ن دیک خو نآلودہون شط چ ا ل ےک ہآ پاک ارشاد 
کرای ہے 'جوخون بہادے اور رک کاٹ دے ا ےکھا "' نے ( اس نر ما کرای سے ) خون بہان ےکی شرط کا ہے۔ 

اور ووسر ےا رات کے یہاں اکر م ڑا ہو خو نآلودہوئے بفیبھی وو علال سے اور اکرش چوا موت خون بھاتا 


: نا بل جبھ_ ج77 کر AER‏ اض شا رک ام ےم 
ضروری ہے اوراگ ری کرک ون کیا اورا سے خو ن یں بہا و ایک گول ہے ےک د٤ط‏ لیس ہے٤‏ اوردوسراتول بے مال 
ے اوردوو ل ٹولوں 1 وج ارک ان 5-1 یل میں رل جن 
اور جب تبرغ کار کے اشن یا ا یکی سن کوک ن اکر اے خو نآلودکرد یا تو علاللی سے و ر ہیں اور بی متلہ مار ے پیا نکردہ 
حش سای تم کردرہاے۔ 
اللغات: 
یف لوار ر یکین ری تر وق 4 ہشت ءگدی۔ بض 4 یڑ ےکی م [مدمی) 
خون آلود۔ یتس 4 رکنا۔ إضیق تی لالمنفذ) لن کا راسن۔ طخلظ 4 کڈ ھا بنں۔ الإدماء ی خرن بہانا۔ 
اھر 4 ببادے۔ افر ی( کاٹ د ے۔ظلف 4 نکمم قر ن یگ 
0 تقدمہ تخریجہ فی کتاب الذبائح. 
کیا شکار کے ر ےکن بنا روری ے؟ 
صورت کل ے کہ ایک : نے شا رکو تر بارا اور تیر نے اسے زک یکردیا اور ای نٹ مکی وچ ہے دہ شکارم کیا5 اگ رزخم 
سے خون لا ہویب نو الا تھاقی شکارعلائلی ےکن اگ م سے خو کٹ بہا تو برای شکا رکی علت اور عدم عات می ںیل سے اور 
اس لے میں نتا ےمتاخ کل فآ راء ہیں _ 
پھلی رائے : چن اتوت حص رات یہاں صرف جن یکرنے سے شکارعلال ہو جا ےگا وام ون کے ےہ کے جا سے 
شا رونا ہو یا بڑا ہو »یوت شکارکی علت کے لیے ذکات ارارک ن ے اور ش یکرو ینا زکا ت اط راری کے دقوع اور ای کے 
تین کے کی ووا او الا ےک جہاں مت ہے ال چک سورا تک ہوتا ے اورا یکی ور جون لٹ 
تایا کی کا رک خن خو ب کاڈ ھا ہوتا ے اورا گاڑ ے نکی وجسے وویں بس مکزا :اس کش جرح بعلت صی رکم ایا 
ہا ےگ اور ادہاء سی خون ببہنااور بہا ناش رکیل موا 
دوسری رائے : اس کے بر فلاف یھو جفرا ت کی راۓ بی ےک عل صید کے لے خون بہہنا شرط ادر رو رک ہے وئ 
صاحپ شریعت حطر ت دنن بھی ادا کی شرط کا ہے چنا ن ایک مون پآ پ کا ارشارکہای ے ”ماانھر الم وافری 
الأوداج فک“ کرد چ رذن کے میں خون باد ے اور رکو ںکوا یی ط رح کاٹ دے اس ےکھا 2ء اس فر ان مق ہک سے 
انہا رد مک شروط دنا ظا ہرد اہر ے الا اتہاایدم کے خر تکار علا ل ہیں ہوگا۔ 
تیسری رائے : وعند بعضھم الخ تار رکا تیس ااگرو وم کے چھوٹا یڈ اہو ئے میں خی لکرم ہے چنا چان صعقرات 
کافرمان ی كام ڑا مونو ڈھارعلال سے خواوخون 3 نہ کل > کوک زم بڑا و ےکی صصورت میس شکار ے خو کا درک 
اش می تون نہ مو ےکی وکل ہے اور جب فکار می خون ی یں ہوگا کیا ناک کک ےک ہاں اکر زم کوٹ مو اور چ رخونع نہ کے 
تخار ملا ل یں ہوگا کوک زم چوٹا ہو ےکی صورت بی خو کا لتا راستہ اورموراں تک ہو ےکی وچ سے موا ای لیے صل 


ر ابلط ہھ ےںوجچھ رس یھ ےار ALES‏ 
صیر کے لیے خون کٹا شط ہوگا۔ 
ولو ذبح الشاة الخ ا کا اگل ہے ےک اض ADE‏ ان اس می سے خاس گلا اس کی بھی حلت 
اور عم عات کے تلق حرا ت متا خرن کے دوقول ہیں 
)١(‏ ابوالتا حم ااصفارے یہاں و ہیک ری ملا لکل ہگ اپار شرط ہے اورووشرط ہا ل معروم ے۔ 
(۴)ابوبراسعاف یٹ کے ہا ںکرکی علال موی کیرک ا کی سما ری رگی سک یں ہیں اور اکر انس میں ذرہ برا ری 
خون ہوت نو رکوں کے کے سے ہہ کر باہرآ چا تاک رکوں کے سے کے باوجودخو کات کنا اس با یکی یل ےکا کرک یس 
خو ن یں ہے پا خون نہ کے ےک ری ماع مکی موی ہ بلح اودارج کے بعد دو علال ہو جات ۓےگی۔ 

صاحب + ا سے ہی سکہان دونو ں تو لو ںکی وچ اٹل لز ری ہے۔ 

و إذا أصاب الح فرمات ہہ ںکہشکارکی نے شکار بر تیرپہھیکا ادر شکار کےکھ یا ا یکی سیگ پا اورخو نآ لودکردیا ا 
شکارعلال ےکا ارخ نآ لو و کی تو شکارعلا ل ناس ہوگاءصاحب افر ہے ہی کرای ج ہے سے ابو لاحم الصظار کے اس 
تو ل کی تا تیر ہوٹی ہے جوبکری یکی عدم ملست کے تق ان سےمنقول ہے ؛کیوکہاعوں نے بھی اس می یلان دمم کیشر کا ہے۔ 
ال واا مى ص لقع عُسْوا ينه کل اي کڈ ولاک شر َال الشاقعی نی کک 
3 مَاتَ الصيد من ء لان اد بذگاق الإضطرًار المَبانْ رالمان م ما گا اه 2 ال اس ب بذگاة ة الإختيار ٤‏ 
بخلافِ مادا لم يَمُبْء له مَابیْن 3 رلا قر" عَليه السام (مَاأبِْنَ 7 ن الي هر مَیث)) ذکر 
الي ملفا نضرف إلى اي عَقْقة َحُكُمَا حُکُما وَالْعَضَو لمن بھہ الصَفَة 7 لا نع علق 
لقیام الْحَيَاةِ فيه ودا حُکُمًا نه رهم سدم بعد هذه الَْرَاحقہ وها اعره الشَرْعٌ حتى لو وَكَمَ في 
الْمَاءِ وَفیه حا بهذو الصََة حرم 7 بین بالا گاة ُنَا حال وَفُوْعہ لم تفم اة ياء اوح فی لاقي 


لی شس شید تج شش ٹہ یو ہش 


ودرےھگ۔ وام 


ان الْمَاَ مِن الي حَقَيقة حَقیْقة رَحَكُما لَايَل امان من الى صَوْرَةُلَاحَکُما بل . 
ترچه ہاے بک جب شر نے شارت ادا تےکر ر کاٹ دی اکا اگل دی لکی وج 
سے یے ہم ما نکر گے ہیں ہلت وضو یی سکھایا جات ےگا امام شای وٹ فر کے ہی ںکہا اک رثکا ران کی دچ سے مرا ےڈ شکاراور 
حضودونو ںکھا ۓ چا یں کے کیک و عضو ز مات اطرا ری کے ذر ہے اک یا کیا سے ءبپنا ید ارد وحض وی علا ل ہوک اور شیا کی 
علال ہوک ےار کات اختیا ری کے ذر یع ( جاور ے ) رہد اکر لیا چا ء برخلاف ا صصورت کے جب ششکار ن مرے ؛کیوللہ ۱ 
( ا ی صصورت میں )عض وکو زکات کے زر ے ال گی سکیا گیا۔ 

مارک دع لآ بقل کا ہی فر مان ےک زنر ہ ہاور ے جو ضذا لن کیا گیا ہو دہ مرداد ےآ پٹ نے مات یکو ذکرفر ایا 


0 ان اہ جلر(م) ڑا کر ےنس .سر اام غار کے پان من 8 
ےلپ اہی فر مان ا یکی کی طرف سوب ہوا جوتقیقا او رحا دوفو ں ط رح کی ہو اور ج عضو چداکیا گیا سے وہای شت پر ہے بیولکمہ 
مبان مت( ہٹس ے ہد اکا گیا ےد تی ہ کوک اس می زگ بای ہے کم ھی دوئی ہے کرای ٹم کے بعدیھی 
اس کا رک سلائت وح ے ای ا لیے شربعت نے اا حیا تک انپا رکیا سے ہا ںک یک اکر وہ شگکار پان گر ہے اور ای مل 
اس طرب کی حیات وام ی 
اورامام شای رو کا یناک اض وکو کات کے ذر سیت چداکیا گیا سے چم ا یکا و 
کے وقت کات وا ع ہیں مول کیرک باقی شکارش رو باقی ہے اورروع کے ز وال کے وقت کے ہو ۓ کے بیس زکا ت نامرک 
بوک یراس میں حیات معدوم ہےءاورتائعبھ یکن سکیا جا سا کیک انفصا کی دج ےترحیت زائل ہو گی ہے ہیکت ضابلہ 
مو رکوہ شکار جو او ریا گی دا ےچرا اکر ووکضوطال وی و گی ہواو رمک گی ہوووعلال کت 
للََاتٌ: 
(i‏ چراگیا ہوا <صہ- وگ الاضطرار 4 اقطراری اور ور کڈ تن 4 ٣ل‏ ہونا می ہوا۔ 
طالافصال ) جرا وا _ احرف چگ 
تیج : 
0© اخرجہ ابوداؤدفی کتاب الاضاحی ہاب رقم: ٢۲ء‏ حدیث رقم: ۲۸۵۸. 
شکار ےکک رلو رہ ہوے وا عضو کا م 
ورت ستل ریہ ےک ای ےت نے شکار پر تیر چیک اور ای تیرنے شک رکاکوئی عض وکات دیا تو شکار پال تان علال ے٠‏ 
وکر یکرم پیا ا گیا ے اور بجی چزعلت کے شر ووی اپا جب عل ت کی شرط بای ی تہ ظاہرےکہ شکارعلالی موگاء ر پا ای 
گض وکا ستل جو اس ےآ سے جدا ہوا ےا بمارے یہا گم ےک دجحضذ کھایا ا جاۓےگاءادرامام شی ھی کے اتیل 
ے اور وہ ے س ےکا اکر ا ںحضو کے کے کی وج سے ارک مرگیا تو شکار او رحضدو وولو ںکھراۓ ہا یں کے یوک اس مض وکو زکا ت 
اطراربی کے ذر لے ای کے کو ے سے اک کی گیا سے لیا طرئ ذکا تی اخقیار یکی صورت میس ال رر سے جدا ہو چاتا 
ےو مبان اور مپان منہ دونوں علال ر سے ہیں ای رح ذکات ارار ی کی صورت میں بھی مہان اور مپان مثہ دولوں علال 
ہوں گے۔ 
ال کے برخلاف اکر شکار نز مر ہے نو ای مورت یں ان کے یہا ں کی عضو مقطو رخ مزا لیس وکا یوک و مضو زکات 
سے مدا ںکیاکیا ہےء اس لیے رٹ پاک ماآبین من الحی فھو میت کو سے و مضوترام اورمردار ہوگا۔ 
نیک وعل: 
ولنا الخ فرماتے ہی ںک عضو مقطو ع کے ترام ہونے پر ہماری دم لآ پک بی ارشاوگرائی ے ماآبین من الحي 
فھو میت اورا عد بث ے وجراستد لال اس طور ے ےکآ پا مطلق الحي زکرفرمایا ے او ی فا 
ےک المطلق إذا اطلق یراد به الفرد الکامل * لع مطلق ]ےعلق بولا جانا ےڈ ای سے فردکائل مراد موتا سے اور ال 


LES ےجو‎ LDL He 
عد یٹ پا ککا مطلب ہے س ےک زندہ جانور سے جوگضوا ل کیا چا تا ہے دوترام ہوتا سے اورصورت مستلہ ٹل غا اورا سے کا ٹکیا‎ 
گضوا ی فت بے > کوت صید کے بدن ےکا گیا شو ایی زندہ انو رکا عضو ے اور مرکا ر یس زندگی تی ے اس لیے وو حقیتا‎ 
کی سے اور چوئکہ ا عضو کےکا ۓ کے بح بھی اس فک رکی سای متو ہے اس لے نھکم بھی اس جس حیات بای سے اورا کی‎ 
سب سے بڑکی دل ىہ ےکش ربعت نے اس حیا کا اتبا رکیاے چنا خی ہاگر بور وض و کے کے بحر وہ انو رای صت پر زندەرہتا‎ 
7 ہے اور یھر یال می سک رکرم جانا ہے ا کی موت بای‎ 

وقوله أبین الخ امام شای و نے ےک کر عضو مقطو ر موعلا ل ٹر اردیا کرو وضو زکات TEE‏ ب 
یہاں ےا یتو لکی ت دیک ہاری ےک ا کض وو کات کے ذر بی الگ ہونے ولا ارد بنا درس تی ے یوک بلس وقت 
وض وچرا ہوا ےا وقت ز کارت تی ہو اس ل ےک ای م کے بع رک بق فگار شس حیات با ہے اور ظا ہر ےکہ 
بقاے 0 کی اور وت بت شیا 7 موک ای وقت صرف ای ے می زکا تن 
ہوگی اورعضومقطوع میں کا ری شق یں ہوگی وفترغ ]ہیر پیل کی میت اورمردہ ہو چکا ہے اورا مل حیات 
معروم ہوگل ہے اور جب حیات معدوم موی ےو پھر کا کے قق ہوگی۔ 

ولاتبعیة الخ ا یکا مکی ہے ےکہ یہاں شکارک تو اورعضو مقطو ر حکوتائع قر ارو ےکرک اس بی حیا ت نیل غا ت 
1 پاک کین ری کے لے اتصال ضروری ہے او رورت لے نل وگ شکار سےمضو چا ہو گیا سےا اتال م ہوکیاء 
بر ایت کا کان تم ہوکیااس لیے اسحوالے ےکی عضو مقطو رم بیس جات شا تن کی جا کو 

فصار الخ صاح پاب فر مات ہی ںکہ بال میس بیا نکردہ جھاری تقر ہے سے یہ بات وا مو یک دہ تار ج رتیت او رجا 
زتره ہواگر ای کےیشن ےک وض وکات لیا گیا تو ود تام سے ادرو ہ شار جریا زتره موک ار زمرہ نے ہو ان کے ن کا کاٹ امیا 
مضوعلال ے۔ 


r وو‎ 7 


وك بان قى في الان من حَياة در مَاَکونْ في الدبو ج ون اة صورتا لاحَکماء ء وَلِھٰذًا لو وَقَع في 


لاء ریه ها ار ليو أو ترڈی من جي أو سي يحرم رح علب سال نول ا فع 
دا أو رجلا ار فخا أو لَه مال قرام أ َر مِنْ ضفي الرس يحرم لمن وجل الان من له 
رکم بء لياو فی قي وأو له يطبن أو فة ال ا5 تر ا لي اجر ر قح طف راي 


Eo‏ کو شس ٹر ور و 4 سے ر تب 


او ار مئه جل المبان رالمان ِنه ل الْمبَانَ منه جي صورة احم اذ ل بوهم بء لحيو بع هذا 


ع 


الجر وَالْحَدِیّْثٌ وَاِن تَتاوَل السَمَك وماابين منه فهر ميٽ الا ان ميه حال بالْحَدِيت الذي رويتاه. 


تنجد: اور وہ ای طر رک میان م یں ہم لوج کے بت زر یات بائی ر ےآ ےکور حیات سے ش کک ٤اک‏ ےار جاور 0 
یا اور کن ان یں ی ۴ یا پھاڑ ما چت سے پلا مک جائے کو دہ ترام یں ہوک اور ای اکل بر مسائل کی 


2 


ول 7- جلر(۴) ای ار کے لیا یر سے ۳ 
232 ی کی ا تھ پال سے 
سے بانس ف “وکا ٹا تو مہا نام ہے اورمپان مدعلا ل »یوک بای می حیات مو ہوم ہے۔ 

اوراگ رکا کر شکار کے دوک ےکردبایا خی نگکڑوں می کاٹ دیا او رکز حص وت ےل ے پا تصف سرکاٹ دیا یا ال . 
سے یاد ہکات د ی ت میا ن کی علال سے اور مان مکی علا ل ہے ای ل ہک مان م رورت گی سے ہک صما ا زم سے 
بعد زنر یکی بقاءسوہوم نیل ہے اور صد بیث کور ا اکرو وگضولوشا ی ےکن بی دومردہ ےا ۴ بھ ل 
کر اکال ےا فڈی ف ن کے وھ روا کا 


اللغاتث: 
اترڈ ی اعرا جب بے پہاڑ۔ سح )چت لقو ائم اھر پائں۔ قد ا ےکرنا العجز4 
کور مک ےک می روصا حت اورأفحیل: 


)ئک یس جو میا ادرعک ما گار کے زندہ مو ےکی با تآ سے بیہال سے اگ کی مز یړ وضاحت ہے جس کا مکی ہے ےک 
اکر ار ے بر نکا عض وکا ے کے بعر شکار س اتی حیات موی ذ کردم چاو رس رتت ہے نو دوصصورجا تو یکہلا سے کا کین جا 
اس ےی ہیل گےء بلاک پہمیت کے اام جار ہوں کے ای لیے اکر اتی حیات دالا شکار پان سار جائے یا پہاڈ یا مت 
سےلڑ ہو کرم ریا سے و دہ علال تی رہ ےگا ءرام کیل ہوگا ہکیونلہ ا کی موت نٹ مکی طرف موب ہوگی ہک پا لکمرنے یا 
۱ ہے ےک رر ا کک ا اس رکا رک علت 
وم تاو انی جانا جاسکتا شلا _ 

اش نے شیا رکا تح کاٹ دیاء یا ا یکاپ رکاٹ دبایا ا لک را کاٹ دگایا رت تل کاٹ دیاءیا 
E‏ ری > یوگ پات چیراورران وره 
کے کے بع کی شکارم حیات باق ہے اور بیحیات نم ا کی حیات سے زیادہ ہے اس لے عام ھی دہ خا ری وکاپ زاو ون 
علال موک کین اس ےکا ایا ضہ ماأبین من الحی فھو میت کے ٹیش نظ رترام ہوگا۔ 

اس کے برغلا ف اگ کی نے کار کے دوک ےکر بے با کے دع سے تصصل ےکا اکر حص کاٹ دباء یا نص ف سر یا اک سے 
زار حص کاٹ دیا تو اس صورت میں عضو مقطو بھی ملل ہوگا اور بای کا ری حلا ل ہوگا ہکیونکہ انس مق ار می کا کے سے شکار 
سور و کی رتا ےکن مرا و ہت وجا ٹا ہے اورشر لیت یل احا م یکا اخقبار ےہ ای لیے اسے مرد وق ارد ری کے اور چوک ہے 
موت جرح سے ہوئی ے اس لیے ششکارعطال بہوگا۔ 
ا سوا لکا جاب: 

والحديث الخ انل و وی سیت ماأبين من الحی الخ "تم" 
بھی داخل ے۔اہزاصورا اور کر ز نرہ رن ےکی جوکخیل دایار وغیر کا عضو مقطو رع اخ رس یضحبیل کےعلال ہے او یی میس اس 


ر مل SEFO O‏ ہے مہی بے (ULES‏ 
ھوانے سے دور دو ریک رمک شاک یں ہے کیو لی ا سکموم سے سی ہے اورا کا مردارعطال سے عد بی اک میس کے 
”احلت لا الميتتان والدمانء أما الميتتان فالسمك والجراد“ ی کے لے دومردار اور دوخون لال ل اور رار 
ا ا O‏ ماأبين من الحى کے موم سے سی و 


عو ے 


وؤ صرب م ابن راسا بول قم رداچ بره بهد الع لاہ اناع ران ضَرَبَةُ من 
قبل القَفَاءِ إن مات قبل قطع ادا - يحل و اس ی ف رار 
تر جم : ری کرک کی گرون بے مارا اود ا کا سرا ل کروی تو علال TT‏ 
کوت خا کک جانا سے اور اگ گند کی طرف سے اسے مارا اگ رگییں کے سے پییلہمرجائے تو صا لیس سے اوراگر نہ 
مرے ہا ت کک ری کٹ انی و عطای ہے۔ 
اللغاث: 
وداج پورکیں۔ انحا ع کرد نکی پک میں سفیدکودہ۔ ب[القفاء پچ پت کدی _ 

اگ رر یکی لور یرون وفع کاٹ دگ: 

مور ستل یہ ےک اکر یت نے جریکیاکردن ری مارک اوراس قد رز ور سے مار یکا یکا سن سے چرا موی ت 
کر یککاکھان تو علال ےہ وتک اوداع بھی موجود سے اوراتہا رد ھ تق ہےت م اس طرں وحٹیا عور بر اے علا کرت اکرو 
ہے »کوت اس صورت میں مفاع ی رو نکی بی یس جوسفید دسا کا موتا ے دہا لکک مم جانا سے اور الی اکنا ش اعت ٹیل 
پند یړ وکا سے۔ 

او راک رگد یکی طرف ےکی جالو رک مارات یرد عا چا ےک وہ ہا رکب مرا سے اکر رگول کے کے سے لے مرا ےت 
مال یں سے »وئ رگوں کے کے ے پیل ذکا ت ن نیس ہوئی ءاپڑا روت بدو کی وا ن ەن 
اکررگیں سرع سد لات سیت د 


ل ات اة 


ولو ضَرَب ما او جلا ولم يبن اِن گان بَوھم الي م رالاند پر ات مل 


سر ارہ زان کو کر ان یرلیہ عر اتر ة لو جود الإبانة مَعْنّى» E‏ 
تید ورای نے کا رکو مارا اورا یکا پاھ یا بی رکاٹ دیا کان اسے دا یں کی تو اکر ا کو ےل جانے اور زتم مندیل 
وا ےکا وم وکن پھر چاو رم ر ہا سے تز ا یک و کیان لال ے٢‏ ای ل ہک یاک کے تا ما اء کے در ہے یں سے اور گر ای 
کے لن ےکا ذ ہم ن و بای طو رکو وکھال سے لڑکا اتی رپا ا کو کے علاوہلوکھانا علال ہے کیو معتا دا کی پا یگئیءاورمعانی دی 
کا اختمارے_۔ 


و انال جلر() SERE SISTER‏ اکا م تکار کے میا نیل ( 


اللغاث: 


E 0‏ وز ہکرت ۔ ب الا لیام با بھرئل جاناہصعمل ہو جانا۔ ڑا لاد E‏ 
العبر تاقار 
تضنح: 
مورت ستل یہ ےک ایت نے طا رکاپ تھے یا ا کا پچ کاٹ دیاغشنکن اسے شکار کے بدن اود سے انی کی گر 
عحضومقطو رخ اس وزان یں وکہااس کے گھرنے اورم کے مت ل ہون ےک نو تح ون پچ رجھی زشم من رکٹ جوا اوراسی لے کے 
یج میں کا رم کیا تو جم س طط رح قمام کا رک کھانا عطال اک ط رع انس کے ا عضو کیان بھی علالی ہے کیو توم ان ما کی وچ 
سے تاو حقبۃتاوہضوشکار ے جرا موا اور نی ماما اہراج عم شکار کے در اخضا کا ہوگا وی اا کا کی ہوک اور شکار کے درا عضاو 
کھانا علا لہ را ے ایر ا1س عضو مقطو ر مکوکی نا کی صلا ل ہوک _ 

إا گر شکا رکا کا ٹا گی اتھ یا یرای پوزیشن میس ہ وک ای کے کھرنے اورم کے مندیل ہو ےک فو م نہ ہو بای و رک وہ 
صرف یکیال اور جلد سے لک ہوا ہو اور پھر شکار مہا کے فو ا سو کے علادہ بای شک رکوکھانا علال ہوگا کیو عضو مقطو ر کے اس 
لوزن میں ہونے ا ا ا ا ے اور یعت میں معا فی بی کا اظتار ہوتا سے لزا کض وکو فار 
ےا نک اور چرا شا کیا جا ےگ اور شکا ری عات ا عضو میں مو نہیں ہوگی_ 


ث ورو Ww‏ وو وو پل و 


قال وَلَایزّگُل صيد المجوسي رالا رالونيء انهم ليسوا م من اَهَل الدكاة على مَابيتاةٌ في ف في الذبائحء 
ولابدمنهًا 727 ابَاحَة اليد بخلاف ب التصراني راليهرديء اهما من اهل الد گاة تار فگذا إضطر ارا . 
زچه: فرماتے ہی ںک ہی مر ادر یت برس ت کا شا رک لکھایا جا ےک یرتک وہ ن کے اا لک میں ہلیم اک کاب الف ا 
مس تم اسے یا نکر کے ہیں ء اور اپاحت صیر کے لیے کات ضروری ہے برقلا ف تصرالی اور وول کے و و رولوں کات 
اغتا ری کے ایل ہیں نے کات اط را ری کے کی امم نہوں گے _ 
اللکَات: 

9ص -۔ إباحت حلت چا ہونا۔ 
تطنح: ۱ 
صورت ستل ہے س ےکرعلت صصید کے لیے ذکات اور ڈ نع ےکن کا تتن ضروری ے اور ریمعت ای سکی طرف ےکن 
ہوں کے جو کات کا ائل ہوگا اور وی٤‏ مرب اور یت برست چوک کات کے ام یں ہیں ای لے ا کا کار کی علا لیس ہہوگاء 
ان کے برغلا فتھرا ی اور یہورئ یکا خارصلا ل اور جات ے »یوک ا نکاذ ج طال ےءلإذاجپ یی اققا ری کے ا٢ی‏ ہیں وذ 
اتراربی کے کی ایل ہوں کے _ 


3 


و نام PION O‏ رر جیب یر اما ارک اش 
گال ومن ری صدا قَاصَابه وم یه ولم خر جه ڪن حيو يتاع رما ار عله هي ويول 
نه هُو الخد وَقَذ قال عَليه السلم ‏ (( الصَیْدلِمَنٰ أَحَد )). 

ترنجد: را نے فا او یت کی کک ی ن تن اکان کے ر اش 
چھردوسرے نے اسے تیر مارا اور مار ڈ الا نو شکار د وکر ےآ ر یکا اورا کے نایا ی جا کا کیہ ورای انت بے ور اور 
آ پک ارشا وکر ای ہے شکا را یکا ےی نے ےچ ڑاے۔ 

اللات: 

لإرمی 4 تر ارا۔ صاب چ ا یلاک الم بغخنه ‏ ا ارقت زی یں لیا احیز متام اہتنا ع مرافصت۔ 
بح 

صور تی ست بہ ‏ ےک ارس ینف نے ھا رکو تی مارااوردہ تی رطا رکو کن اسے زیادہ فی ںآ اور وہ ہی اس مدکی و 
سے شک رات یقت اور براقت 2 پڑاء برای ٹیس زندگیبھی موجود ے اوردق افو کک ن e‏ میں دور ےآ ری 
نے اسے تی رسے ما رکم ہلا کرد یا تو ش راج تکافیصملہ ہے س کشا د دوس ےآ و یکا ہے یوت ای نے ا کا کا تما مک ا ہے اورحد یٹ 
ش سے الصیذ لمن اخ ذکےں نے شکار رقاب پیا شکار کی ا یکا سے اورا شکارکوکھا بھی علا سے روہ دو ےی نے 
تکار ہو ےکی عالت میں اسے مارا ےئنس سے کات اقطراریی اق ہو کا سے اورعلت صی ر کے لے زک ات ار یکی ے۔ 


و ےر ا ہے تو رھ لایس سے لے وا وو 3 ا و کو وا رھ تھے وہ سرن 
وان كان الأول اَثْحَنة فَرَمَاه الثاني قله للاول» ولم یوکل لاحتمال الموتِ بالثانی وهو لیس بذکاؤ 
ا PT‏ الا گر سے اپ 0ہ ٠ْ‏ ا e‏ ای ا ا روو پر د9 IG‏ 
للقدرة على ذكاة الام حتیارء بخلاف الوّجہ الاولء وهذا إذا كان الرمی الأول بخال ينجو منه الصیدء لانه 
اس سر تی ص ا سے سو سے ا ۳ ا س‫ ۳ 

ےل وو کے وو وت ھا سا او کہ 9 کی ہے 7ک 7ے ہس وص و چ دو ۴ رد .د 
حینئدذ یکو ن الم ت مضافا الى ١٠‏ الغانےء اما اذا کان الاہ ل بخال لا منه الصید بان لایبقے فيه 
د یکون لمو الى لرمي رت - ل 2 ل یسلم ۾ 7 بن یبھی ری 
2 ھن ت و ٗ۔8ے ٹیا 5 کے 2وو ص کے ر 0 ل ا2ے تو 932۵ 5٤‏ ك 
من الحياة الا بقدره ماييقی ي المذبوح» کُمَا اذا ابان راسه یحلء لان المموت لایضاف الى الرمي الثاِنيء 
ےی جو و ور و و ا اک 


لان وجو وَعَدمَة بمتزلة 

رچه: اوران ENE AE EEE‏ ین سک ےکن اس ےکھایا 
4 جا گوگ دوسرے کے تیر سے مور کا اخال سے اور دوسرا تل ذکا ت نہیں ہے کوت ذکات اختیاریی پاثدرت ے 
برغلا ف کی ورت کےء اور م اس ونت ے جب کی تیر اندانزکی ال عال یش م وک ای سے ششکرپ ےگا کو اس وقت شکار 
گی موت دوس ری تیراندازیکی طرف موب موی کان جب کی تی ندازئی ال مال می وک ای سے کار واش ر ےگا 
ای طورکہ اس می اتن بی حیات اتی موی نہ ہوں میں ہا رہق ہے تھے ا کا سرجداکردیا ہو شکارعلاللی ہے کیو رموت دوس ری 
ر کی طرفو بک ہے اس لی کا لکاوجوداورعدم باب ہے۔ 


ر ال RL‏ سج n‏ 
اللات: 

ٹانخنڈپہ ا س کا خوب خون بہایا۔ ار ماه ا کو تیر مارا وذ کاۃ ذعء طا ل/ن۔ یجو ہہ جاتا ے۔ 
لبان پ4 چداگردیا۔ ۱ 
ووشگاری کے بعد دیجرے شڑکار زی 7 

صورت لہ یہ ےک ہار پیل دانے تیر ا تراز نے شا راو مارکر ا ےت یف یکرو اوراس میں راقص کی قوت اور طاشت 
کر وی مم ندل 1 ھن ما ی با ہس رور ی بھی اس برا کیا اور وہ گیا تو صورت ستل یس پرکورہ شکار 
پیل س فک بوک مکی کے داسے می اندا زک ملوک ہوگا لکن ا ےکھانا علا نیل ہوگا یرتک ا یکی موت می ہے اتال ہ کہ دہ 
و ا ہے عالائکہ دو سے کا حم ہکرا اس کے س کا ہیں 0.8" 
لے سے اس جانورییش رافص کی توم ہوچگی ےلو اب ای کے تن میس کات اغتیا ری ن ہے اور ذکامت اقتا ری ترت 
ہے انف ری سے ما کک ان کے انارک کل فر ن کان ا یریت اور نے 
کی قوت مو جود ہے اس لیے اس ےکن میس کات اط رارکی صن ے اور دو ر ےکا ملا یکی ملت مل مث ہہوگا۔ 
ایک وضاحت: 

وهذا الخ فراے E‏ لایو کل کا یل کہ ہکوہ کار کےکھا ےک ونور رار دیا ے وہ 
ال ورت ٹل سے جب پہلا تبرال رح اکم رک فار نرہ ی سکتا ہواورا سکی حیات توح ہو اہر کرای صورت میں ای 
کی موت دوس ری رٹ یکی طرف سوب موی بن اکر پہلا تی راس ازن می لگا ہ ھکاس سے شا ری مو کا ال کان ہو او راس 
کی زندگی کاکوگی یں نہ ہو بای طورکہاس میس اتی حیات جو یک ظط مو چا نور یں رک سے ا ہاو رکا مرن سے اک کرد ہوا 
دو علال وء ای ل کاب ا کی مو کودوسرے می کی طر ف و بن ںکیاجاث ےگا اور ا یکا ہہونا یا نہ ہونا بہار ےء اور جب 
موت دوسرے ترک طرف شوب یں موی فو ظاہر ےکا کی نبت سرت لے وارکی طرف 7 اور لے وار کے ونت 
چگ دہ جانورشکارتھاءاوداس یں صید یت بات ی شی ای لے ودعلا ل ہوگا کیک کات اط رار ی قان ہوچکی ہے۔ 


٤ی‏ ردا 


ورن گان لی اول بال ویش من اید ر ات فی ونو ن اة كر کا کون الج بان 


کا ن تيش يرما و دوت على قول ابي سف تما حرم بالرمي الثاني لن هذا القَذُرَ مِنَ الْحَية 


4 


لع عر با عت مہ کو لی بحرم 3ع ها ادر یز اليه مقر عند کب 


3 


جع 95 رر 0 


هبه قَصَارَ الوب ف وَالْجَوَابُ فيم 3ا كان اول بحال يَسْلَم مه الصَیْد سَوَاء وَلَاتَحل, 


نا : اوراک بی تیراندازی اس عال شش م وک ای سے شکار زندہ ہر وکن eT‏ 
حیات سے زیادہ ہو ال ریت رک دہ ایک دن ما ال ےگ زد رو تا ہو امام ابو لوس یھی کےقول بر وہ شکاردوسرکی تیر انرا زی 


7 ہے ہلر) AEA DIHE‏ اکا م کار کے ات 
ہے تا میس ہوگا ۵۶ 9 ہہ اکوئی اتپا یں ہے اور امام مجر رڈ یہ کے بیہاں رام موا اس لی ےکن 
کے مہا ند یکی اس مقت دا رکا اختبار ہے جیا کا نکا بی رہب مروف سے بابزا ا اعم اور اس ور تکام جب ہی تیراندای 
اںعال ٹیس وگال سے شکار بی عتا ہو براجہ ہے اورا رعلا ل کیں ہوگا۔ 
اللَاتُ: 

یعیش پچ ند ہر بنا مد فال ر می پچ تی یکنا 
ایام الو اوسف اور ابام رکا اخلا ف: ۱ 

صورت ستل ہے س کاک شک رکو یہلا تی راتا تت لگا ہوک ا کے می ےک یکوئی امیر نہ ہوت جم اس میں بھی اتی حیات ہا م کے 
دوحیات ون کرو چالور ے زیادہ موشل انل لے کے بعددہ ایک یا نصف دن زندہ ر ہکا موت امام ابو پوسف وش ہے ہاں ایی 
حا ت کو اختبا یں موی اور ڈکا رک مو کو سے تم کی طرق ملسو بک کے اے لال قرار دیا جا کا اور دو ہے پر اور 
دوسرے وار سے کا رکی علت اوی اش کی ہوگاء ای کے برخلاف ایام کہ شیر اش وزے نہاں کہ اس در ےکی حیا ت کی مجر ہے 

اس یی ان کے بیہاں کا رک موت میں ری خا نی کے کل وق ل کا ا ال موک اس لیے ری خی کی دجے دہ ششک رام ہوگا۔ 

صاحب بداہیذر ماتے ہی ںک۔اماممعجھ واھ کے یہاں جوم سور منلہ میں سے می مر صی رکا و یحم اس صورت می کی 
وک جب ,ہلا ہے ےڈ نت یہا ں موی حیات 

کا اتقپار ےا مرا سے ز یاد ہیا تکا لبر رچ اوی اختبار ہوگا- 


ردت روا 


g9 yT‏ 2ص جم ار ا ا o1‏ گے پل علد کک تم 
ال الاي ضاین ریہ لال عراصت جراتاء ران يالرشي اتلف صدا مَملو کا ل انه مله 


و 


بالرّمي المفخن وَهُو موص بجراعیہء وَقيمة املف تحبر يوم الإتلافي. 
رجه فرماتے ہی کہ دوسا اتی رانداز پل کے لیے شیا ری تمت کا ضا ہوگا علادہ ال بء کے سے پیل شکار کے وار نے 
نتصان بيا سے کیک دوسر ےش ے رک E E‏ وچسے ہاش 
ارا لک و کا تی ادرشکار سمش کے نم ے کیب دار ہدیا سے او دحل کی تمت اتلاف کے د نکی مت موی _ 
اللغاث: 
اكت ضا وس E‏ کی کروی ے۔ 

ووسرےشکا ری عمانآ نے کی صورت : 

مورت متلہ یہ ےک ہاگ پیل تا رک نے شکار برا تات تم ےکی تک شکارکی طا ت وقوت سلب ہوی یھی اور وہ ضز اتتا ' 
سے نار ہو کا ناء اس کے بعد دوسرے نے اس پ کیا اور ای کے لے بی شکار ہاں کنن وکیا تو اب دوسرے شکار ی بر شکارکی 
تک مان واجب وک جو وہ لے شک ر کور ےگا کوک ل ری وا رک کے ا کا با کک ہو چکا ہے تا یم دوسرے شک ری 4 


Hy‏ میم یھی SRL‏ عععاشس 
پر ےئ ام ری مک ن ات وه بل یہ کے جلے کے بعد شکارجس ہوزیشن میں تھا اوراس وقت ا کی ج ہت ہی 
وی دوسرے غکاری بر داجب ہوگیء یہاں ہے بات کی ذ جن یش ر ےک یں دن شکار ہلا کیا گیا ہے ای د نکی تمت دوسرے 
شکاری برو اجب ہوگی لیم ادامکی تمت اس پر واج بجی ہوگی ؛ چنا اکر بوم احلا فکوا کی مالیت پان سو(۵۰۰ )گی ء اور پیم اداء 
کو چو سو( ۷۰۰ )وی لو دوسرے شکارکی بے با و( ۵۰۰ )تی واجب ہوں گے۔ 

ل اه اريه 5 عم أ َل حَصل بالني بن گان الول بال يجو أن يسم الصَيد من الثاني 


7 ووا سو سر میم سر ہر 


بخال لايَسْلم ا الصَید 4 ِنه ليكون لقنل كله مُضَاا إلى الثاني وقد قتل خیوانا مَملوکا لول مَنقَوصا 
بالْحْرَاحَة قا يمه كملا گا دا قل عدا مَرِیٔضء وَاِنْ عَم أن اموت حَصَلِ مِنَ الْجَرَاحَتيْنِ أوْلَایُدری 
ات e‏ 


کچ صاحب برا فر ہا سے ہیں ا لکی تا بے ہے ےک جب ری معلوم ہوجائے کیٹ دوسرے تیر سے ہواے بای طورکہ پپہلا تیر 
اس حال میں لگا ہوٹس سے غار کے یی ےکا امکان ہواور دوس راس حال میں لگا ہوٹس سے کار کا ہوا الہ ورال دوسرےجر 
کی طرف شوب ہہواس حال سکہاس نے ایا انا کیا سے جود وسر ےک موک تھا اورزغ مکی وج سے متیدب وکیا ھا ءلر ادوس 
لے تدا نک ضا یں ہوا کے اس سورت میں جب کی بارتلا مو لکیاہو۔ 

اوراگر ہہ بات معلوم وچا ےک موت دولوں زتموں سے وا موی ے پا علوم ہو کے ( کون ی۵2 
سے )فو زیادات میں فر ماک دو سرا ای چ رکا ضا کن ہوگا سے اس کے زم نے تقصان جیا سے پچ رشکا رکی تہ تکا اس حال کے 
سات ضا ن وکاک وہ دو زول کے سا تھے روب ہو یرای کےگوشش کی نصف ت کا ضا کن موا _ 
اللغأث: 
یلم جا ےگا مقو ص ہہ :اکل کملا) پر ے کے پیز ےلو پ۔ 
نان وا ست ل مر لقصل : 

اف ابا ہس کہ ال میں دوسرے شکاری رجب ضا ن 6 جوم او رتل ہیا نکیاگیا ے و ملق ہیں ے٠‏ 
پگ اس میں یھی ل ے اورووٹخصیمل ہی کہ یہاں و جرب عمان کے جوانے ےئل نی نیس ہیں۔ ۱ 

(١)ے‏ بات دا ہو جا ۓےکہشکاردوسرے تیرانداز کے لے سے مراے۔ 

)٣(‏ یا لوم ہو ہا جک شکاردونول کےکھلوں ے مراے۔ 

(۳) یا یتلوم ہو ہک کی کے گل سے مر ےا ب اکر کی یکل ہوکشنی رلوم ہو چان ےک شکار دوسرے شیا رکی کے 
لے سے مرا ہےء باطو کہ پیل کے لے کے بعداس کے م رجا ےکا امکا ن قوی ہو اب ووسرا ارک اس کا ری تہ تکا ا 


ر۰ أ + RULES BPR SOY OS‏ 
بوک سام فا رک قب ت کا ضام نیس ہوگاء بل یوب اورنشم زدہ شکارکی تم ت کا اہن ہوک کیو اس نے ای ط رع کا 
شکار ہلا ککیا ےہا یں ط ررح یار غلا مک کر نے سے بی فلا مکی تمت واجب مون ہے اک ط ررح زی اورم یوب شکار مار نے 
سے یوب ت یکی تمت واجب موی _ 

اوراگر دوسریی یا تی ری کل ہولج یمعلوم ہوک شکار وولواں کےتملوں سے مرا ے اکس کے جملے سے مرا سے ا ںکاضلم زہ 
ہو کے و ان ضورثوں میس زیادات س زاود امام مجر ویو کی صراحت ےا دوسرے شکاری بشن ان واج نہوں گے 
(ا )ن نقتصان (٣)ضمان‏ نصف تمت (۳) قبسم کے نص فک مان ۔آپ ایک مثال سے اسےککتہچ سام شکادکی ری 
تمت خلا سو(۰۰٠)‏ رد پأحیاء پیل شکادکی نے اسے ڑش یکا تو ا کی تمت پا و(۵۰۰) ری اور جب دوسرے نے اسے ڑ یکی ت 
ا لکی تمت اد (۰۰ہ) ر ی فو وتک دوسرے کے لے سے غا رک تمت می سو( ٠٠٥‏ )روھ یی کی ہے اس لیے ضا نقصان 
کے طور برای پر سو ( )رو ےو اجب ہوں گے؛صاح پاب نے یضمن الغانی مانقصتہ جراحته ے ا یو یا نکیا ے۔ 

اب دوول E‏ وج ے شکارکی موی مت ( ج بلک )یجن رد (٭٠٠روپے‏ می دوس )۳۰٣(‏ رو گی 
آگئی اورا کی بالی تک کر چا رس ( ٠٠‏ ) روپ ےکی د کی دوسرے شکاری پراس تھ صف سین دوس )٥۰٢(‏ رو ے واجب 
ہوں گے ا یکوصامپ براے نے ثم یضمن نصف قیمته مجر وحا بجر احتین ے با نکیا ےا کے بعد دیھا جا ےک 
ان احوال کے بعد شکار ےوش تک یکیا تت ے؟ اگ رگوشت لا دوسو(۰۰) رو ےکی تم تک ہو دوسرے شکارئی بر ال کا کی : 
صف ن ٭(١٠۱)‏ روے واج موں گے ےے صاب ناب ے ثم يضمن نصف قيمة لحمه ے یا نگیا ے اور رام 
۱ ر ,1 

Kr 5‏ ےھ ےر کی پا کک 


پ- ہہ ہے ا اور ے2573 ۶ر کا تس کا ہے کو ا ا 
اما الول انه جرح حَیوانا مملو کا للغير وَكَدنقَصَة فَيْضمن مَانَقصَة اولاء وام الثاني فَِلانَ المَوْت حَصَل 


ا سر دو ۶گ د ےی رھ ع مد بر رھ 9ے ہے دود ڈ دےھو 003 
بالجَرَاحَتینِ فیکون هو متلفا نصفه وهو مَملوك لغيره فَیضمَن نصف قيمَته مُجروحا بالجرحَتینِء لان 
بے ہے ےو و2 ےا حر ےچک ہی 2 رھک وی کب ک2 کی کد کک ےم ے 
الاولی ماكانت بصنعهء والفانبة ضينها مَرة فلايَضمن ثانياء اما الثالث فلان بالرمي الأول صَار بخال 
م ا ےل ےر ادس روھ س2 بے یو و رر رمو در کو درگ رر رو 
يحل بدگاۃ الإختيار لولا رمى الثاني فهذا بالرمي‌الفانى افسَدَ عَليهِ نصف الحم فيضمنه» ولايضمَن 
ED‏ کے ہے ٤‏ م سے لئے ت سے ۶ھ د ,3 
النصف الاخرلانه ضمنه مَرة فَدَحَل ضمان الحم فيه. 
کا : ر پہلاضان ت دہ ای لیے اجب کاک نے دوصرے کے لوک فیا رکو زگ یکر کے اس می س پی راک دیا سے پا 
لے اس چ کا نان د گا ے ال نے ”یو بکیا ۱د بادوسرالما ن او وہ ای وج سے واجب ےک موت دونوںل زو ںکی وج ے 
اجب ہوگی ہے اذا دوسرا اس کار کے نص کو ضا کر نے دالا ہوگا عالائہ وہ تکار دوصر ےکا مملوک ے پرا دوس اشس برو 
ارا یں کا ری نصف قب تکا ضا کن ہوگا ءکیونکہ پہلا نم ال ک ےکر نے سے کل ہے اور دوس رہے ز مکی دہ ایک م رحب ضا ہو چک 
ہےابذراددبارد ا کا شال نکی ہوگا- ۱ 

رپا ترا عا ن نو وہ ال وجرے داجب ےک شکار پیل تیر سے اس حال بی تھا کہ وہ کات ایا ری سے علال ہو جاتا اکر 


۶7 ہے جلر۵) SS DDE OX‏ اام ففکا ز کے پان یش ٤‏ 
دو نس اسے تی رق اا لیکن ووسر ےی نے وو رات اتر e‏ اس لے وہ اس لص فکا ضا ہوک 
کنن فآ زک ا موک وتک ایک مرح دو ا یکا ان دے کا ے اورا ان یں کوش تک مان ال ہو چکا ے۔ 
نکد نت ےکی ولیل اورت قو جے: 

اکن میں دوسری او رتس ری شکل میس دوسرے غا رک پر جو تین عمان داجب کے کے ہیں یہاں سے ا کی دعل میا نکی 
ہارتی ےکا عاصل ہے س کہ پہلا شی نھان نقصا کا وجوب ال دچ سے و ہے مل وک شیا کو زی 
کک کے اس می عیب اورت پیا کان ی "وم" چوک وہ ٹکار دوو i‏ 
سے مرا ا ے اور سض مار سیرہ 17ھ پہجروں پا جرا م شا رک صف 3 مت واجب موی اور زم ویره 
کاکوئی ہشما نکی واجب ہوگاء کیرک ان نتصان وہ ادا ءکہ کا ے اور اس ھان کے تخت مک بھی جاوان دقل ہے اس لیے الگ 
سے اس پان ن رئیش واجب ہوگا۔ 

او رضا نئال لیے واجب ےک 027 کی ترادا زی کے بحر وہ شکار ای ازس یش ت اک اسے ذکات اخقیارگی کے 
زر بے علا لکرلیا پا کر وصرۓخی نے ترما رک اسے پلا کچھ کروی اورا کے وش اوی ام کردا 7ر 
شکارکی نمف بت داجب ے ای ط رع ال کےگوش کی کی نصف تست واجب ہوگی اور دوسرے صف کی تمت واج ب نیل 
9,00 ټم تکوواج پکرالازمآ را وی ا مک ا 
ادا کہ کا ہے ای لیے اب اک بر صرف نص ف داع دک تمت ی داجب موی _ 
وَانْ گان رمَا الول ن َالْجَوَابٌ في حُکم لابََة کر فما اا گان الرامی غَيْرَةُء وَبَصِيْرُ كُمَا إِذا 


ر 2 ر ہے اس کے وور 


بل فاٹخنه ٹم ر رما انیا انر لايح لن الثاني محرّم دا هدا 
تھے : اوراگر یتش نے جی ششکارکودوبارہ تیر مارا 3 اباحت کمک جواب اس جوا بکی طرحع سے جو اس سورت میس سے 
جب تیرانداز یل ےکا شی ہو اور مالسا ہو چا ۓگا یس اس نے با ڑکی جو نی ہی شا رکو تی مارا او رکا ری ضرب لگائی بردو سے نے 
اسے تار ر ےکآ وال کن ےکک دوا ارام کے دالا ہےءاییے ہی پک حم ے۔ ٠‏ 
اللغاث: ْ 

طاقلة جبل )پہاڈک چدل۔ اٹخۂ) ا لوخت ز کرد ۔ 
دو مرا تراماد سے شیا رکا 1 

صورت ستل ہے ےکی ط رع دوس رفس نے تیر مارنے سے شکارقرام ہوجاتا ہے اک طرع اگ ایک مرج ینس نے 
شکار مارکر اسے کردا پھر دوپارہ اک نے خیر برک اسے کروی تو بھی وہ خارصلا لیس ہوگا یوک لے جلے کے بعد کات 
تیا ری سے وہ غا ری علا ل چک تھا کن دو ہار تی رچلک ای نے اسےہقرا مکرد یا ءا یکی مشا لوں س ےک ایک٢‏ نے پھاڑی 
چون پر ٹیم ہوۓ غا رکو با دک رخ زئ کردا اور پھردوپارہ اسے تیر مارک ہلا کروی اور ےکر اوی تو شک رعلا ل کی بہوگا کیل 


9 اناپ © رسھ ۳ ام ما یش _ م 


دوبارہ ذکا رت تیر یکی روتک مالک اتی نے کات اترا ر یکواتچا م دیا ے اپا یط ررح اس صورت می شک رام 


ےا یط رح صور ت مسنلہمی بھی فا رام موا _ 
قال ویجوز اصطياد ميو گل لحم مِنَ الْحَيوّان وَمَالایزکل لاطلاق ماتلونًا والصید لايختص ا 


سس رر ے 9وو ر E‏ 


سس وع :(( صيد الملوك رانب وَتعَالبُ > و کت می ابال )) ولان ضيه 
نتقاع بجلدہ و شعره و ریښه أولاسْيِدقا شره ر وکل ذلك مشروع۔ وَالله غلم بالصّوّاب 
ر چہ: نے ہ سک کول الم اورغی )کول اللھ توا نکا کا رکرنا ہام ہے ؛کیونکہ جما ری حلادتکرددآی ملق سے اورا 
کول ام جیوان کے ساتھ ناکد ہے کین وانے ن ےکہا ہے بادشاہو یکا شکار و اورلوعڑیاں ہیں بئان جب میں سوار ہوتا 
ہوں تو می راشکار ج رات مند با رلوک ہو سے ہیں ء اور ای سل ےک خی ر کول الم مکا شکار ا سک یکھال یا ای کے بال یا ال کے بے سے 
فاد و جاک یکر ےکا سیب ہے ی ای کے ت رودو رک ن ےکا سبب سے اوران ل سے ہرایگ ام رمشم روغ ے۔ 
ارتب نرک تعاب )ی بت لوسری۔ فا ریشب شعر 4ب ل۔ استدفا ع € دورکرناءبنا۔ 

شکار صرف لال چانوروں کے ساتھ ناک یں ہے: 

ورت ستل ہے ےک جم سط رع ماکول ام چاو رو ںکا غار علا اورساحع ہے ای ط رح خی کول ام انو رو کا شارت 
عطال اورعباحع ہے ؛کیونگ یق رآ نکری مکی ہیآ یت ”و إذا حللعم فاصطادو “ی ے؛اوراس میں کول الم اور خی الول ام 
کیکوئی تیر ایس فعل یں ہے ای الا طلاق ہرط رح کے اند رکا شکارعلال ہوگا۔ 

اسعل لل دوسرکی وکل ہے ےک افناصیدگی ول م حیوانات جا نان ین ے٠‏ بی حوانوں کے علاودانماوں 
ہی ا سکااطلاق ٢را‏ ے چتاچہ واذا رکبت فصیدی الأبطال مٹ ابطاِ سے بہادرم دمراد ہیں اوران پصی رکا اطلاٹی ہوا ے- 

مدان خی )کول م کے کار کے جوا زیی وکل ےس کاک چران کےگوشت سے انھکیس ہوتاء تا پم ا نک یکھال ‏ 
ان کے پال اوران کے بو رہ سے اتغاں ہوتاے یا رکا رک کے ما رکرانے سے ان کے ش سے تفاظن سے لاس جوانے 
ےکی یر کول !عم میدانو ںکاضکار درست اور اکر 


444 


7 ا ْا بل چلر() SLA E OX‏ 95 رن او رکروکی کے احا وسال 5 


31 2 ران او رگم وی کے ا کام وم ائل 6 


صا کاب نے ال سے بم تاب الصی کو ییا نکیا ہے ادراب بیہاں ےکا ب الک کو ہیا نکرد سے ہیں الع دونو ںکو 
کے بعد وکر ے میا کر کی دجہیہ ہ ہکان شیل سے م رای مل ما لکا ماج حبب ےا م را کے بالتقائل صی رک فت 
عاماورتامم ہے ال لی تاب الصی دک کناب ال رہن سے پیل ہیا نکیا گیا سے۔ ۱ 

ران کے لغوی اورش گی معن خو ركاب ٹن مرکو ہے جوعبارت ےت تآپ کے سا سے1 ا 
ارهن لَه حيس العَيءِ باي سب گاء وفي الشَرِيكَة حمل الشَیٰء موسا بحي بهن يقاو مي 

و ت و ہھہ ود6 سو ص رم ہ وأ کوو ر4 رار و ص ی د بر 9 

ارهن گالدیون رَه مشرو ع لقوله تعالی رمان مقبوضة4 (سورة البقرةۃ:۲۸۳) وَلِمَا 9 0 عليه السلام 
(( إشتوی من مَهُوديٍ ِعامًا وَرََنَ بها رة )) ود انق على ذلك اَوجُمَاع وه عَفَد وق إجانب 
اموق فر اتی رف ازب وهي لکنا 
رچه: اى رکو ںکمرن کا نام دنین ے خواہ وہس یبھی سیپ سے وہ اورش رات سای چ رکا ےن 
بے یں کو ںکرن ٹن کی ضول با یل رن ےکن ہو یی ٹرۓ, وز مغ تح ہے: ا ےک ارشاد خداوندی گت 
”فرھان مقبو ضة“ ادرال وج سےگھیمش روغ ےک ہآ پک ان مر وی ےک ہآ پ نے ایک ببددی سے فلغ یدااوراس 
کے کٹ میس اپٹی ددع اس کے پا کروی رع یاء اور رہن کے جواز بر اما بھی مضعقد ہو چ ےہ اوراس لک یکر صولی یکی 
جانب کے لیے رن ایک پت عقا ےا اے جااب وچو کیک رتاس کیا ےک اورو وی القالدے۔ 
لایس پچ ردکناء بن رکرنا۔ وا شَاء 4 صو لکن پر الوا ے لینا۔ ور ع 4 رہ ڈو یق ی ی کے لیے 


afin OES 
 _یراوم کیا چا دالا گل ۔ الگفالة شات اور‎ 
.۲۳۸۵ اخرجہ البخاری فی کتاب الاستقراض باب من اشتری بالدینء حدیث رقم:‎ 0 
: ر کے لی اورش گی ی‎ 

صاحب کاب نے ا عبارت شش رن کے لوی اورش ری کن جلا ے ہے ال ار لے اس ےو تکوخابہ کیا سے ۔ 

چنا چ فر سے ہی سک رین کے لوی ن ہیں ”حبس الشی“ اک چ کور وکنا ترآ نکر مل ے ”کل نفس ہما 
کسبت رهینة“ یج سے سے ہویۓ مکی کے سب گوں ہوگی۔ ۱ 

ران کے ری اوراصطلا یں ”جعل الشی محبوسا بحق یمکن استیفاؤہ من الرھن یئ ین قرش ویر 
0 کک و ں کرت کرای کے ریت عق نکی صولیا ین اور سای ہوجاۓ- 

O‏ رئ کا جو ت کاب اللد سے ہق رآ نکر مکی ا ںآیت مل ے ”وان کنتم علی سفر ولم تجدوا کاتبا فرھان 

“a‏ ضة“ كرام سز س مو اور ری وره لین ےکی نو بت آ جاۓ اوردتتاو ہز کے لم ےکوی کا تب ہم دست نہ ہو (فرضش کے 
9 اون چ زک کہ ای برق کراواور چوک سفرمیں میعمو] ای طر کی عالت ی آنی ے ای لیے علی سف رک قر 
ری گی ے وسراو رت رد دونوں مل رن وار 

0 عدیٹ ےر نک وت بای طور ےکآ بک نے ایک بیہودئی سے ف یرااوراں کے پا ای در رشن رکودی۔ 

0 اجار سے ا کا جوت ا طرئ کہ لو ری امت اس کے جواز اورانعقاد شن ا 

O‏ تاک سے ا ں کا کت لول ےکن طر کنات مس چک شک یکی طرف ےل ہو ماج ے تکفا تکی 
وب ےش فو لکی رصولیالی میس بای ہوپائی ہے اورمکخول مہ پاسالی محا لکر لیت ہے اک طرح ترش می ں بھی رئ نکی وج سے 
وصول یگی ماب خد ہو جا ی ہے اور مان سای رام نکوشرشل دے دعا ے اور چون کال رو اور چا ر سے اس ران 


ےت 
3 وو کون ر- ر تاو as Ov‏ ہن 7ئ۳ ہے ت 
ال الرَّهٰنْ ينعد باليْجَاب وَالْقولِ وم بالقبضء ا لي کات برد ئا عق ٠‏ 


الع اة وَالصَتکةہ ابص شَرْط اللْرَوْم علی ما ِن شَاء الله تقالى» وال مالك ماه يرم 
2 ۔ پ رس 


الْعَقَدء رلانه بِالمَال ٠‏ الجا فصا ر گال ¢ لن عفد رشق فَأَشْبَة الْكفَالَگ ولا ماتلو نا۵ 
ب خت س انجاہیں فضار ل رپ و 


والمصة ر الکفرون خرف الْقَاءِ ۽ في مَعَلِ الْجَرَاءِ يراد به ه الأمرء ولانة عَقَدٌ برع لما أن الرَامِنَ 


Ir 


لَایَسَتو جب ابه على الْمرْتهنِ شَيْتَّا وَلهٰدا ابْخْبَر علیہ قاب مِنْ اِمُضَایہ ما في الوَصِيّة وَذِِكَ 


ALA EDE 0 جلر(م)‎ 022 0 


اض ثم يفي لہ الله في اہر لوان قب بحي عفر محرو ع قاب ا 
ھا : فرماتے ہی ںکرران یجاب ول سے عقر ہت ہے اورت ےمام ہوا ےلج مشا رک نے فما اک ری نکا 7 
ایجیاب سے کیک دہ مقر ہے ترما سے پدا ہو چا ۓےگا تھے بی رادرصدقہواور قیفر دی شرط ہے جیا کان شا ءاش تال ۱ 
جھماسے جیا نک یل گے۔ ْ 

امام ما تک دلو یڈ ماتے ہی لک ئو عق ے لازم ہد جانا ے یئگ ید جا بین سے بال کے تیر ہے لپا کی 
طر ہ وکیا اوراں لی ےک بسو یکا عقر ہت کالہ کے مشاہ ہے از ول وہآیت ےج فک کے روز سور 
جرف فا سے ما ہوا ہوا ےکی جزاء یش امرمرا ادوا ہے٤‏ او رای ل کہ رن ایک خت تر 200 ور 
یش مرٹین یی چک تی وی لے پروی کیاہاے ازا نک رۂ ضردری ہے کیے میت م چ اوراز 
کہ ناڈ کے ذ ر بے ہوگا۔ 

را زرل روا یہ کے مطاقی فیعض م لیے بے اکنفاءکرلیا جات ےگا شض ےت ےت 
قب جج کے مشاہ ے۔ 


اللََاتٌ: 

<- جرد لی صرفل 000 اش کا رانیم د دالا مود 
جار یکرنا۔ فالخل یہ ومون کل چو دیناء درمیان مل ما تہونا۔ 
رہن کے عق ر ہو نے کے ل: ۱ 

ورت صل یہ س ےکہ ہمارے اباب وقول سے رک کے لیے رک ہے اور قضہ ا سکیا شرط ےی ران اور ران کے 
اچاب وول سے رین نع ہو جاۓےگا اود جب یم رہن پ مرن ہک لیگ و رن ام اویل ہوا ےک ال کے پرخلاف 
تی مشائ ن لاعلا م نواپ رذ ادرفم رست میں ےکچ ہیں عرف ایججاب تی را کا رک ے :تول رک یں ےا نک 
ر بی ست ھک ردک عق رر سے اور عق تر تر سےقول ول سے ورا ہو جانا سے اوراس کے قول کر شر یں ہوناء 
اہزا ران کے ےکی قو ل کر بھی ش یں ہوگا ٠ے‏ جبہاورصدقہ عق تر میں او رتا جرع کےکلام ن ارجاب سے د سے 
ہوجاتے ہیں ءاسی طرں ان حرا ت کے لیے قیض ر۲ نکی امیت کے لش رطیس سے بک عق ران E‏ 
نض رط ے۔ 

وقال مالك راء ٤‏ الخ اب امام ما لک وٹ کی پاک ہے دوفرماتے ہی ںکررئن اییاب وقبول سے منعنق بھی ہوگا اور 
لازم بھی ہو چا ۓگا اور ای کے لیے زیر شر کال ہے ہکیونکہ رن می اند ی را ان اورم نکی طرف ے مال ہوتا ےاپزا 
ال مھ الے ے کن کے مشاب ہے ادد ےل دم کے نی اض شر ااال ہے ء اس س لوم رن کے نی بھی قفش ریس ہوگا۔ 

مز ران میں ڈگ عفد ادس تاس ال ہے مارک امت کے لے تشر یں سے ابذارکن 


لم ال جلرز(ع) E RL TS‏ 
۱ کی قمامیت کے بھی دض شر یں ہوگا۔ 

ولنا الخ فرماتے ہی کہ تہ کے قمامیت را کے ےمش روط ہونے پر ہماری بجی وکل ق رآ نکر مکی ہے سیت سے 
”فرهان مقبوضة“ٴ ' اورا یآ یت سے ان لال الس طور ہے ےک اٹہ تی نے رہ لوقبو ہو ےکی وف کے ات لے 
ا ج اف 2 ا ت22 وک 20 
کے پک ایی ران کے لیے لا زم اورشرو رک ے۔ 

دوسرکی دل ہے س کد پان مصدر ے اور ای بے فا داشل ے اور یکل ج ڑا کی ہے او رف فا ء لگا ہوا مص در ج کل 
اء م ہوتا اذ وہ ام کے ن میس موتا اپا ”فر ھان مقبو ضة“ کن ہوگا اس حال یش ر٠‏ کا موا لک وکا پر جح کی 
کر کر وتاک رہ نکائل او رل ہوجاۓ ء قح شرط ہو ےکی ایک وکل پک س کردا قق تر ہے کیونکہ جن کو رام نکو 
عون ےلو نیا سںلتقی اور تھی رام نکورئن کے لیے جبورکیا چاسکنا ےکن مجن کے تت وصولیا یکو پت دکر نے کے لیے رم 
کا نغماز مرو رک ے کے دمت ایک جر ے اور کی 27 ضولبالی کے لیے اس کا نغاذضرورگی ہے اور را ای ولت پائڑ 
ھا جا ےگا جب اس بپ حرج نکاقض ہوک اس لے اس جوانے ےکی اتام رہن کے لیے اس پر فضمش روط ہونا یوم ہوتا 2 

ثم یکتفی الخ 0/0 ی ر 
تیک الفاط وک رتیت ےکک کرای را کن پر لازم اورزوم سے یی ظا ہرالردا کا صل ے اگ عق د سش روغ ک ےک مک زف سے 
اور یں اس وصف مین عق ررد کمک ت ہونے میس ہم قرع ہم کر سج تج 
ایے میگ یلیہ سے تام ہو جات ۓگا۔ 


رر و9 ےو 4 ورو 


عاتب بے e‏ نش 


بخلاف الشرَاءء له اقل للضمَان من الا الى المشترى ولیس به بمو جب ياء وال اضخ. 


زچه: :امام ال ولوت وٹ سے متقول ےکر قول ل کے بغت خاک ہوگا یوک خص بکی ط ر کی ایت راء 
ا نکوواج بک نے دالا ےہ ب ظا ف شراء کے یوت وہ با سے مشت ر یکی ہاب ا نل کرجا سے اور اہتزاء داجب کی کرت اور 
ول اول اع سک 
مون ہے ر قض ےک صورت: 

بے دات امام ابو لوف ولچ ے قول ےکا کل ہے س ےک اکرش مرمون ازٹیل منقول مونو اس م کیہ ے قیضہ 
تق نہیں ہوک برای کے بوت اورکنں سے لتقل کرنا اور مر مو ن کوم رہن کے جوا ےکر نا رط موگاء ای ےک قبضے ر٦‏ 
اتاء دجو ب ان کے و انے سے قب صب کے در ے میس سے اورقری صب می اق لکرم ش شرط ہا لے قبضہ رن میں 
کیش وا تال شط ہوگا۔ 


7 نال جلرؤرم) ۱ کہ تیب نے ALN‏ کک رین اورکردیی کے امام ئل جا 
بخلاف الشراء الخ ا ے برغلا ف شرا وال تسد ال رہ را یکو قا سکرنا و سے کیونکشراء میں 

می کو ہاگ کی طرف سے شت ر یکی ط ری لکن وتا ے اورشراءابتراء موجب ما نپھیییس ہےء اس لیے ان جوالوں سے شراء اور 

رن رق سے اود ایک دوسرے قا کا وت ن نے اکن تاب راک ٹا وم ںظاہرا روا سیکا تبص ل اورفو گی بی درست 

ےاورقبض رن می ق کان ا مرمون اتیل قو لات ہو افر قو لات _ 


ا r‏ فص ڈوو ورود I2 uf G29‏ رور و 


قال فَإِذا فبصَۂ المرتهن ہے مو رو رر و سو ود رت 


۳ 


لاهن لار ان شَاة مَلَمَ ون اء رَجَعٌ تی اهن ِا ٤‏ ذکرناہ 


لایحصل قبل . 

تتجد: ر ہے ی کک یر جب مان نے رون بے کر ل ای عال سکیم شدہ ہدہ خالی ہو او شیر موو شی مون 

تقد رک تام ہو جا ےک وتک ہکا ی تعض پا لیا گی لہا عق لا زم مو جات ےگ ادر ج بتک مرن را پر قبضہ کر ے ال وق کک 
رائ نکواخیار ے اکر چا ےا ا کور ا اکر چا ےا رہ سے اع راخ کر ے ایس ول کی وچس ج د ہیں اہ 

روم د شع سے وکا ے 022 ل تصورما ل یں و 


اللَات٘: 
م حورا کد ہکیاہواء ہر اکیا موا قرغا فار E‏ 


نض کے لخ رر ین لا زم میں ہوتا: 

مور ستل ریہ س ےکہ جب ر٤‏ ن ی ون ٣“‏ ت00 شال سیک اراک شر داور وم 
مفرغ موی شی مرن را ر سامان ت مواور و شی کی موی مرہون کےساتھ پی رای طور پکوئی چ ہوگی نہ ہو کے 
ران ررش کک ہین اس پر خی رمرمو آم گے ہوں ٠‏ رمال مرن از شع ین 0 پا ںو رت نکائل اورگسل 
ہوجا ۓگ اور تا م ہو ن ےکی وج سے عقر ران لازم ہوجا ےگ الہٹد جب کک مر نشی مرہون پر نی کر ےگا ای وت 
کک رام نکواختیار ہوک اکر دہ چا ےو رمو نکومٹن کے جوا ےکردے او راک چا ہے جن سے اع راخ سک نے ؛کیونک کم چپ ی ہے 
عون کر کے ہی ںکہ اض سے عقر رن لام ہوتا ے اور کک قصو وی ع سے ہی ماگل ہوتا ہےء اس لیے ت سے جل پیل 
رن می اع ا اودارا فک گنی اش ہے۔ 


نال واا ا ف طز ف کم ران اک ا مر 
الین بھاکہ لوہ لہ امام لاہن ال 


وور 2وو 55 رکچ r‏ 9 2 یدھ ور 


لايَصٍیْر مَضمُونا بالين» رذن الرَّهُنَ وة بالڈیٰن بَا کہ لَابسقط الڈینُ عار بهلاك الصكء وها 


م 
GES‏ او 
۾ ! 


ن اللزوم بالْمبْض اذ ذ الْمَقَصَوْدُ 


9 ا ر2 


7 س٥‏ 
ن قالها ٹلاٹاء لصاح غنمه غنم وَعَليه غرم قال وَمَعتاه 


و کٹ ایا جیلرم) کڈ ج2ت یناو کرد امام کل و 


اص و ےو 


لان بعد الوثيقّة يداد معتی الصِيّانه» وَالمَقوُط هك بصا مااقتضاه الَقدء اذا لَحق بصیر بعرض 
الك رَهَوَ صد الصََانَة. 
تزچه: فرماتے ہی ںک جب را جن نے شی رمو کون کے ر دکردیا تو وو رہن کے لوان س رٹل وچا ےک اام شاق 
ٹڈ فرماتے ہی سکع ہون کن کے فیعض ٹس ابات سے اور ای کے بلاک ہونے سے دین میں سے پھ کی سا فیس ہوک کوک 
آ پا نے فر مایا رن ن نیس ہوگا آپ نے اسے تین مرتبارشھادف ایا فر اب کے صاحب ران کے لیے ال یکی عت ے اور 
اک ےا ںکا جوا نی ہے ف مات ہی کہا کا مطلب ہے ےک رین دی نکی وج ہے مو نکیل بہوگاء اور ال ل ےکہ رڈ رض کل 
مفبڑٹھی سپا ای کے پلاک ہونے سے دی یں ساط ہوگادستاوی کی ہل اکت پیا لکرتے ہے اور رای وج سے ےک یکی 
کے بعد میات کسی بڑھ جاتے ہیں اور بلاک تکی وج ےق رش کا سقو ط متا سے عقر کے مناٹی سے »کوت سو مدکی و س ےن 
“عو ہلاکت مل ہو جات ےگا ج بک بلاکت میا تک ضد ے۔ 
اللَات: ۰ ) 
إل يعلق )4 نہ پانرعا جاۓء تہ روا جاے۔ غنم ناکد ناغرم وانءذمہ دارکی ان ولیس _ 

و ٹیڈ گی منائت۔ الك )تادید ریک نوت ۔ 
0 اخرجہ دارقطنی فی سننہ فی کتاب البیوع؛ حدیث رقم: ۲۸۹۷. 
اوراا شمافچی ووک الا ف: 

مورت ستل ہے س کہ جب مین ی مرون پر ےک ووم چزاں کے یمان میں واقل ہوچا EE‏ یہاں 
مر کا مرہون پر جو تہ ے و و قیضۂ مان سے شی اگ رم ون پل اک ہو چا سے و مو نکا ومن اس ےت دان م سا قط ہوہاے 
گا اس کے برغلاف امام شاق لھڈ مرن کے تی ےکوقیضۃ امامت مات ہیں اورشی مرون کے ہلاگ ہونے سے من کے دی 
سے ایگ ری بھی اق ایی ہونے دی ء اور اس سللے می ں کپ کے اس فر ما کرای سے امت لا لک ے ہی ںکہ ”لایغلق 
الرہھن ملصاحبہ غنم وعلیہ غرم“ ن رہ کون کیا جاۓ رہ نکی تفع ت کی صاحب رہن یکی سے اوراس نقصا نکی 
اکا کے ف سے ہے٠‏ ال حدیث سے امام شاق ول کاوجراستدلال بوں ےک جب کطافظوں میس وعلیہ غرہہ کے نر مان سے 
رن اورم مو نکا تقصان اورجادان راہن هی پر لاز مکیاگیا ےا ظاہر س ہکم ہو نکی ہل اکت سے دی نکا سقو عفر مان دی کے 
شوم ومطلب کے فلاف سے ج ررر ست یں ے۔ 

اورا سک ےک ی ی بل یت رع دی نکی مضبوٹ او ریک بب اورڈ رجہ ہے اور ہردہ جو دبک کی کا زر ہے ہو 
ال کے ہلاگ ہو نے سے دن اس ہوتا ےت رض کے یکی جانے وای وتوہ کی ی دی ن کا زر کیہ ہو ےکن اس 


7 لہا لر ` 1ط REE‏ سسعت سمل ۲ 
کے ہلاگ ہونے سے د من سا ڈنیل ہوتاء ا کی طرح سورت ستل ںی شی مرہون کے جلاک ہونے سے دن سا یں مو 

7 دوسری صا یث یہ ےک عقد رن سے دن مس ہنی پرا ۴ا ے اوراں سے قا قت وصیاعت کے مہم 
ومطل بکوقو بی ت تی سے اب اکر ہل اکس رمو نکی جفیاد پر دی کو سا قر ار دیا جا فے ظاہ رہ کہ ےکن کے مفتضاء اورطشاء کے 
خلاف ہوگا اورسقو پا وی نکی صو رت شی مرن نکا تن منرت پل رک شی ہو چا ےکا اپ رای جوالے ےکی ہل اکت رمو نکی وج سے 
عدم قوط دی کا قائل ونا بی بتر ہے_ 


ر 2 ر ووو رر و سو وی" 2 اي ٤ےہ‏ 9 f A‏ سے 
وَلَتَا وله“ عليه السلام للمرتهن بَمْد مَاتقَقَ قرس الرهُن عِنْدَه ذهب حَقَكَء قله عَليه السلدم ردا 
Sl ©‏ صر ص EE‏ رکو ب سے ہج وی و عم و و ہے ھ 7۸۶4ی 7ھ 
عى الرهن فهو بِمَافیء مَعْناه على مَاقالوا إا اشبَهَب قَيمَة الرَّهْنِ بعد مَا هَلَكَء وَاِجْمَاع الصحَابة وَالتابعینَ 


على أ الّهْنَ مَسْمُوْنٌ مع اخياافهم في يفيه قافول امائ حرق له وَالمْرَادُ قله عليه السّلام 
لیلق اش على مَاقالوا الاحَتبَاس اللي بان يَصیر ملو گا له گڏا دُگر الگرخی عن السَلّف. 
تن : ہماری دعل مرن کے پاس رگ نکاگھوڑابلاک ہونے کے بعد ال س ےآ پاک فر ان ے ”ذهب حقك“ تا 
ت ہوکیا او رآ پک راك ےک جب رن تب ہو ہا ےو وہ اس کے مت کل ہوگا نس کے ےن 0ق او کی 
صراحت کے مطا لبق ای کے ن ہیں جب ران کے بلاک ہو نے کے بعد اس کی قبت شتی ہوجاۓ ء او رمیا وتا تین رشموان الد 
ا کا اک بات پراجماعغ ےکر راون ہوتا ہے باو جد بک ہکیفی تی عضمان مم ا کا اختلاف ہے ءلہنا ابام تکا ڈال موتا اما 
کی مال یکرم ہے۔ ۱ : 

ارآ پک ےر مان ”لایغلق الرھن“ سے اعتبا کی مراد جیا کہ مشار نے فر مایا ہے بای طو دک دنن مرن 
کموک ہو جاۓ )اما مک ری نے تعضریات ماف سے ا سے ی میا نکیا سے۔ 
اللقاٹ:--- 

فق 4 ہوا ضا ا بلاک ہدنا۔ یی پچ اندرھا ہوناء بے دضاحت موا سورت مال وا دمو بانا۔ ا شتبَة ) 

شت مون گے ہونا۔ واخ رق ) پھاڑ نالف تک نا۔ فلا یغاچ دروکا جاۓ۔ 
9 اخرجہ ابن ابی شیبۃ فی مصنفہ فی کتاب البیوع باب فی الرجل يرهن الرهن» حدیث رقم: ۲۴۳۲۳۳۔ 
9 اخرجہ دارقطنی فی سننہ فی کتاب او وت رقم: ۲۸۹۵. ۱ 
احا فک طرف سے اپ موقف پر جن دلا اورامام افق ہٹوک جواب: 

رن کے ون ہونے رصاح کناب نے اتا فک طرف سے مین ری چ ر ای ہیں : 


0 عد یف مش ےک ایک نحص کے پاس رم نکاکھوڑابلاک وکیا تھا نپ نے اس ےر مایا تھا ”ذہب حقك“ 
ترا م موک ی جب تم نے شی مہو نکو ہلا کروی و انس کو می ہار جو بین تھا کی ت وکیا اس سے ہے باک کر 
ساس ےآ کٹ کمن مون پاللد گن ہوتا ے۔ 

O ۰‏ یل س ہہ صد یٹ ے ”اذا عمی الرھن فهر بمافیہ“'سشقی جب ری نکی تہ ت مشتبہ ہو جا ۓکی اور ا ت 
ہکوہ ورین کے برابہ سے با ای س ےکم یا یادہ ےڈ ای سورت یش رن ادرو ین دوٹو کو بابرا دک ہی کے اور اگرشی رول 
لاگ ہو چا کے تو دی ن ھی سا قط اور پلاک ہو جات ےگا ءا ےکی علوم ہوا ےک رک مون ہالد بن ہوا ے۔ 

O‏ ترک وکل بی ےکر رہن کے مون ہونے بر رات کیا او رتاک اجا سے لیا رک نکوقبض“ اام تکہنا اما 
کی نالف کر نا ے اوراجما کی تخالفت ہا یں سے۔ 

والمراد بقولہ الخ صاحب برایے اہم شالق وی کی یی کر رہ مد ی لاان کا جواب د ےے ہہونے فر ماتے می ںکہ ای 
حد یٹ کا وو مطل بیس ے جوایا مم خاک وی نے مھا ےہ بلک ا کا جع مطلب ےس ےک ھرٹجن کے لے پور یی مہو ن کا با کک 
ہون درس کن ےہ ہاں اما وکا س ےک گرم رمو نکوفر وخ کر کے مرک کا قر ض ادا کیا ہا سے اور اک میں سے چ جاتے فھھو 
لصاحب الرھن سن وہ صاحپ رن نکاے اور اکر چم بڑ جاۓ فعلیہ غرمھ ی صاحب ران کو وہ بر کے د بنا ہوگاء ال 
و اب ا ای ی ل ا 
ت سا اون وو ان ےہ و سو ہے تہ ری 2 چا ا 71 کے 
ولان القابت للمرتهن يد الإستَيفاء وهو ملك الد اخس »لان الرَهَنَ يني عَن الْحَیْس الذائمء قَال الله 
“٣۳ص۴‏ و ےد ر رر ر I‏ ے ي 7وو دق ر ر رد نے سے ے ل رو 
تعالی کل نفس بمَا كسبت رهينة#ه (سورة المدثر: ۸ وال الهم شِعر:((وقارقتك برَهُن لفاك له بوم 
تو یں a 9 I9‏ ےس و ےی لااو A A‏ و کم کی یکا 
الوداع فامصلی الرهن قد عَلَقَا))ء والأحكام الشرعية تَنعَطفٌ عَلی الالقاظ على وَفق الانبَاء ولان الرَّنَ 
د و و EE‏ کت 3 ہت ہد r‏ 2 2 ےه رس 2و 7 5 
رة لجانب الإسيفاء وهو أن َون مُوصِلة اله ذلك ابت بل الد وَالحَبٔس ليقع الم مِنَ الجْحود 
ماق جحو ارهن ارهن َون عاجرا تن نفا ع به فارع إلى قَصَاء الذي اجه أو جره . 
ار :ورای کمن کے لے وصولیا ۴ ت خابت ے اور وہ تم اون سکی ایت سے کیو رک کسی وا یکی تر وجا 
ہے ال تھالی فرماتے میں پر ان اۓ اعمال کے بد ےکوی سے او رکیے وال کہا ر ا ےو کل ای رن کے اتر 
تھ سے جداہواہہوں ی کے لیے ری کے دن پارا کدی ےل رک کو ہوگیا اور اک شرع بر د ےۓ کے موان ی الغا ہے 
ای ٢و‏ سے ںاور ای لک یک رن وصولیا یکی ہاب کے ےم بی می بای طو رک بی مضبٹھی وصولیال ی تک بانے وای سے 
اور ے چچڑ ملک یړ اور ملک ی سے ثایت موی اکا گار سے ان جو جائۓ کین کا رن کا ر کے خوف ے اور کے 
ران مرہون کے قا ۰ ناجھ اک 7 ") رین یس جلد یکرے۔ 


1 لیے جلر(م) جا تمہ سر LAER‏ رک اورکروئی کے ایام وای 
اللات: 
الا ختَاس ی رکناء بتر ہونا۔ االاستیفاء کیہ اورا !اص٥‏ لکناء بصو لکرنا۔ الد ہہ پات مہ وا الحجس کہ روکنا۔ 
یی نجرد نا ء تلا نا۔ الام کہ بیش ر بے دالا۔ رین کول ءقید۔ و فکاگ بی چوناء بدا ہو نطف 4 مال مون 
جھکنا۔ الحو د 4اا رکرنا۔ ماق اند یہ ڈر۔ یسار ع جلد یکا الجر گی جیوری۔ 
رک نک تصوراورا کا 14 فا رو: 
صورت ستل ےسک رشن کے ڈر بی مرن ن کان اور ا کا اخحققاقی ینت ہو اتا سے اور دہ با سای راک سے اپنا قر ق 
وصو ل کر لیا سے یرتک رک نکی وجہ سے مر نکووضصولیال یکا م حاصل ہو جا جا ے اور ای تی کو من ید اور مک شس ےج رکیا جا 
ےک مرہون پر ھن نکا زی ہوتا ہے اور وہ اسے اپپنے پاش دو ےکی رتا سے٤‏ اور یراس وجہ سے ےک رہ نا کن ہی 
روکنا ہے خو رآ نکر کم نے اسے ا یسن می استعا لکیا ہے ارشاد غداوندی ے ”کل نفس بماکسبت رھینة“ک ل 
اپ اتھالی بدکی وج ہے گہوں ہوگاد کے یہا ںی رہینة مرھونة “ی محبوسة ے۔ 
ای ط رع کلام انشد کے علاو لام الزاس می بھی رہ نجوس بی کے میس ے چنا مہ شار کے ا شر وفارقتك برهن 
الخ سیر ناس کے مع میں سے او رشع رکا مطاب ہے ہہ کک دن سے میں کے سے جا ہوا ہوں اک دن سے مرا مال ہے سے 
ک میراد تر سے پا یکیو ہے اورا ہکا مرش رع ٹیل الفاظہ کے افو معا ۶ط ہو ے ہیں ای لی ےک جب از رو ۓ لقت رہن یں 
ےی میس ےآ ازو کے شر کی بیس می کے کن میس ہوگا۔ 
ولان الرھن الخ ا لکا ماگل ہہ ےک رک دی نکی وضو یکا ایک کہ اور پقت ر لہ سے یرتک درن کی وج سے ران 
مرن ےت رک۱ ارک ںک رکا ای ےراس یدش ےک گر س قر ا ایکا رکرو کا تو مرن رگ نکا کا کر ےکا او ری 
اا وا کا مہو نکی 2 ا سے مات مہو نآھد ی کا زرو مون ےر ران کے ہو تے ہہوئۓ ران 
کل ن ن و ت کے قیضے میں ای کے پا یھو موی ےک چچوکلہ راہ وا ی رورت رک سے 
اورا کا ول اک میں لگار ہتا ہے اس لیے دہ جل ات جر قرش ادا کر ےکی لر میس کا د بنا ےکر ض ادا مک ےی رمو نوا سے 
نے میس نے لےء ای ےا کہا جا تا ےکم دنن جاب وصو لکا وشت ہوتا ے۔ 


گی کے ے بیں ب22 3ت و ور تا تر ر 1 کں, 15 دے دی ےو و 2 4 ر و سب 
وإذا كان كذلك يبت الاستیفاء من وج وقد تفرر بالهلاك فلو استوفاہ ٹانیا يودي إلى الربواء بخلافِ 
الد اقا کس رھ 7 2 00س اس ےت چ سس تہ بح رت ےر و ہے و دہ و ۶ بی 
حالة القيامءلانه ينقض هذا الإستيفاء بالرد على الراهنِ فلایتکررء ولا وجه إلى استيفاء الباقي بدونہء لانه 
ہےہءے 2٤‏ 

لابتصور. 

هو : 0 7 7 72 

رح چه: اور جب ورت مال ہے ہے کن وج روصو لک نا خابت م وکیا اور ہل اکت کی وجہ سے بوصو کر پنت وکیا اب اگردوپارہ 


مرن وصو لکرتا ہے نے تی الی اکر بدا ہوگاء برخلاف رک موجوور سے ےکی حالت کے ای می ہک راک ودای کر نے ے وصولیالی 


( اک اہاے جلیڑع) و رڈ رر nl AREER‏ اکا سال جا 
شم ہو جا ےکی توصو ل کر ) کرر یں ہوگاء اور ع کے بقیر با یکووصو لک ےک یکو سور ت نیس ےہ یوگ تو ر یں سےا 
رن کر شض راۓ د ن بر بک گونہ قش ے: 

ال سے پیل را کے م٢ن‏ کے پا کول ہو ےلو جو ملک دادور مک میس ےج رکیا ہے اوراے جاپ ولا ی کے 
وشت راردا ے چا ھال اس ےک وجراستیفاء یج راردے در ہے میں اور غاب تکررے ہی ںی رول 0 فض اور 
من دجراستیفاء سے او راگ رش مرب بلاک وما ےلو اسے اس ملل جا ےگ ہڈا ی رہن کے پلاک ہو ےکی صورت 
یس مرکین ےر من سے مر پر گول گرا درست یں ےاورا ارورقول ارتا ےلو وداور رپا کی طن ندم بڈھاتاے۔ 

امت اکرش عرہون پلاک نہ ہو بکلہ ہا او رمو جو واو رمن اسے راج یکووایک کرد ےت اس عصورت ٹیش اس کے لے انا 
تی یی انا قرش وصو لک ےکا ہے ؛کروکمہ جب وہ رائ لوا ی کی چ زد ےک ت ظا ہر کہ راک سے اپتی چیز لگا اور اس 
صورت میل شی مرہون پر قیٹ اور 1 وچ ہے جصولیا یکر یں ہوگی > وک حطر دائ کا بال من کے پاس تھا ای طرح 
مر نکامای رائ ے ا تھا ین دن ایی ص99 

ولاوجہ الخ بیہاں سے سوا مقدرکا جواب دیا گیا ےء سوال ہے س ےکی ھرمون کے ہلاگ ہونے کے بعد تر کی 
وصولیال کوآپ نے ربا قرا دیا ے ج بک ایک صصورت اک س ےک مرج نکا راہ سے دوبار قرش وصو لکنا رپا د مو سکی 
00 ا و سو روا لگ :بزاان ٤اک‏ تل 7 
مون اورمل رق بای سے اور چون ملک یر اورمل رقبردوفوں ری نکامقائل یں ءال ےم مون کے پلاک ہو نے رات 7 
س می ہیا yy‏ امن ران سے مکل رق وضو لکرتا ےا یہد ہا یں موک 

الاب رت ان مات ات را تک و کل ن -س-.' 
!خر مک رق تور یں ےلپ زا اکر مکل رت ہکی وصولیا یکو جائزقراردے دیاجائے مل یری وکیا ی کارا رلا ز مآ ےک جو 
مفضی الی الر با ہوگاء ای لے مک روصو لکر ےک یکول صورت نیل ے۔ 


د دس ے 7 کی دےوو ٤ے‏ 


رَالإسعيفَاء يَقَع بالْمَاليّةہ اما اين امان حتى كانت عة ُن علی الرَاهن في حاتم وگفنه بعد ابه 


سرپ وو یرد و رش ٹوو۔ و ي ہد مَانة قايوب عَنْ ق 


رگا قيض الرهنِ انوب عن 4 فض الشرَاءِ إا اشتراه المرتهنء أن العَيْنَ ما ب عن قبض 

روو ےد دھع۔ رر کا ا 1ا 1 5 
صان َالِ َوب ت تد اساب رهلا بح لته وان سر ےت 
فی الْحَرَالّة. 


تنجد: اوروصولیالی مالیت کے ذ ر بے ہوگی ٢‏ ر ہاش۳ ن تو دہ ابام ےئ یکم رمو نک ف ٹا لک حیات میں دائمن کے ے موک 
اورا کے مرنے کے بعد ا سک اکف کی (رائمن ہی کے ڈے ہوگا) ترز تہ درک ن قب شرا ءکی اہ یں کیک جب رہن نے 
ری نکوخر لیا کون بین رن بات ہے لپا قب ابات قبضہ ضا نکی نیا تک کر ےگا اورحتقیہ رک نکا مو جب وصول فی کے 


7 031 جلرزم) SF OX,‏ ےر جیب چک رن اوک دی کے ا ھا وہ سال چا 
ت ےکا نبوت ے ادر ہےحناظہی دی وای کرت ے ہر ا کی ضردر یات یل سے سے چجلیا کہ 
جوا ٹل وتا ے۔ 


الات : ‫ ۱ 
ما4 تت مالیت۔ وا لاڈ پچ حا تک رن فو اکن _ 
ذرکورہ پالات رے پر ایک اشکال اور ا یکا جواب: 

عبار کی ایک سوال مقر رکا واب ہے سوال ہے س ےکم رمو ا دن ساقس ہوا 
چا سے ئگ م ہو ن کین لا غلا م کو اورسا مان ے اور درن رو پیے چیہ سے لپنراد بین اورم ہون یں انس یس ے او رمچانست 
کے فی نکی وصولیال کک نکد بہت مرمو نکی ہلاکت کے بع رک یکویا مرن نے اپنا ن وسو لی کیا سء ای لیے اسے ال 
کان ملنا جا ئۓ ؟ 

ا یکا جو اب دےے ۸ے صا بکماب قرا کے ہی کور ستل ل مرن منک مالیت سے اپ کے وصو لرل 
سے اود مالیت کے جو الے سے درن اور جن میں مانست موجود ہے ء ای لے اے کر اقترا کنا درس کال ہے۔ 

رہ تین مرمو کا فو ین مرہون مرن کے تہ میس امامت موتا ہے ای لیے اگ رین مرہون غلام دظیرہ موتو ا کی 
زت ٹیش رائکن بی پر ا کا لفق واجب ہہوتا سے اور اس کے هر نے کے بعد رات بی اس ک ےکن وش کا انا مکرتا ےک کے 
ات مو ےکی ایک وکل یکی س کاک مرا ی م رمو نکوخر یر لے تو اسے شراء کے ے ددبارہ ت کنا پڑےگاء اس ی 
Op‏ 2 پہلا بضغا دہ قب ایا ت تھا اور بض شراء ے اورقیض شرام مون ہونتا ےا لیے مر نکودو ارہ فی کر نا موگاء 
TT‏ بجی بات اا ف س کین ان مرن کے پا امات ہوتا ہے اور وہ ای شا نکی مالیت سے انا وصول 
کر ہے۔ 


1 ام ای لی کی ول شل جواب: 

وموجب العقد الخ صاصب ہرای نے اس عیارت سے امام شای یہ کی دی لعف یکا جواب دیا ےکر چوک صاب 7 
بہت دب یس سوکر اش ہیں اور امام شاق ول کی دمل کی کے بت ےگ ر کی ہے اس لے ہآ پک بوت کے لے اس بھی یہاں 
یا نکیا جار ےت تک جوا یم دشرا ری د ہوا شی نے عق را نکا مو جب رظ قہ بل مین بای تھا ء*صاحب ہدابیڈر ماے 
ہہ کہا ے مو تب ق رار دینا درس کیل ے» مک عقر را کا اور ی موجب ہے سب ےکہال کے ذر بے مرج کو وضصولیالی رہ 
عاصل ہوجاۓ ادر ہے سقو یا دی نکا سب ب یں ہے جیما کہ امام شای وای نے مھا ہےہ بک ای سے د yT‏ 
مون ہے اور رائ خواوکتیا بھی جود اورت خر مور رہ نکی وچ ے وہ مر کان اواءگر نے بور ہوچاتا ہے اوراگر اتان سے 
رمو مان کے پال پلاگ وما ہے نے چوتگہ اس پلا کت سی 6 وصول ہوچات ےل لا زی طور پر رائ یک کی : 
ذ فار ہو جاتا سء اود بی یجوالہکی طرع ےک طرںح حوالہییش جب تال علیہ ےد ہن واجب ہوتا ہل لاز ا لکا مہ فار 


و ناب جلر(۴) BEERS PETER‏ کروی کے اظکام ومسائل 


وجات ہے ای رع بیہا بھی ہے۔ 

راپ ۶ ٤ي‏ 7ے وص وودر د کی ےک کو وت و عو کو کرت رتو 

قالعاصٍل أن عندنا حكم الرَهْنٍ صيرورة الرّهْن مَحْتِسًا بيه باثبّاتِ يد الإسيَيفاءِ عَليه وَعِندَۂ تعلق 
د و تو رد 7 - 7 پ9 ۔ رر ڈو سے 7 تب 

اڈ بِالْعَیْنِ اسْيقَاء من عَينا ايع e‏ الأصلين عِدّة من الْمَسائل المختلفِ فيها بين 

وبيتة عَدَدْنَاهًا فى كفاية المنتهى جملة منها أن الراهن مَمَو نوع عن اوسرد ڌاو للانَقاع, انه يوت مو موجه 


تر ور ر ر 


وهو لحاس عَلَی الذُوَامٍ وَعنْدَة لایمتع من هن لَتافي مرجب وهو تعينة للع سان ایق 
في أا الْمَسَابل إِنْ شَاء الله تََالی. 


رچه: : او حاصل کلام ہے ےکہ ہمادے بیہال ہکا م ىہ س ےکم من نون کے قرٹ ےک موس موتا ے اور اس مراک 
تبش جصولیالی ابت ہوتا ہے اورامام شای وی کے یہاں ری نکاعکم جصولیال یکی خوش سے درک کی سےا ہون چ اور ہے 
وتسول با یئن سے ین کے ذ رہہ ہوگی ء اوران دوٰوں اسلو پہ بہت سے مسا یک جا 7 ا کے درا یا ن لف 
یہ ہیں اود ہم نے ان س بک وسیل کے سا تج ےکنا انی شس جیا نکردیا ے؛آھی و سے ایک ستل ہے س ےک راک نکش ون 
وائیں ص۶ 28 سے روکا جات ےگا کیرک بر مب رشن کے فلاف ہے اور وو مو جب اعتبا کي دائم سے اورامام شالق 
لٹ کے بیہاصں راہ نکوا یکا م کیل دروکا جات گا کیہ ہے وجب عق رک کے متا کیل ے اور وہ مو جب مہو نکا کی کے 
لیے ن ونا ہے اور باق ج تات مال کے دوران انشا ءاب رآ پ کے سا سن ےآ میں گے۔ 
اللغاث: 

صر وة ہ۲ جانء برل جانا۔ الاسر 5اد 4 اونا تقو بْب فو کر اء ضا کرنا۔ الب اقیٰ 4 ب ماندہ۔ 
اخا فا تکا پنیا وی کر : 

صاحب ہراب خلا کلام کے لود پر یغرم سے ہی ں کہ مال میں مارک بیا نکر د ترمو کا حاصل اورخلاصہ ےس ےک جار سے 
پال د مرن کے د مین کے بد نے می کول ہہوتا ہے اورا پم نکوید استیڈا من وصولیا کا ت مکل ہوم ہے اوراہام شاق 
بھی کے یہاں د کا یں ین رہن کے ساتھ ہوتاے اورممنجن مہو کور وخ کر کے این ہن وصمو لکرتا ےج را رے اور اام 
شای ویٹ می کے ان وار 8۶ 7 ہہ ہہ ہے شی اذ ہا نکی خاطر 
۵ ۸ ")ھ9 ےک 
فروخ تکرنا چا ےو ہمارے بیہاں اسے میق کی ے کیو ںکہ ای اکرنا عق رن کے موجنب می اعقب ی دائم دا کن 8 
خلاف ہے اور ظا ہر ےک ہموحب غق رکا مک رن ندرا جن کے لیے درست سے اور نہ ھی ھن کے لیے ء اس کے برخلاف امام شاق وی 
کے یہاں راج نکواسترداوم ہو کان مال ہے اور اسے ا یکا م سے یی سکیا جا ےگا کیرک ابام شای ولیہ کے یہاں عقر 
را نکا مو ج بی مرہو نک ی کے لیے تین ہونا سے اور درا جن کے استزداد سے ا تین میں وغل لیس ہوگا :اس لیے اسے بین 


7 ابا جلر(م) 6 70 یج سور 7 رین اورگروٹی کے اکم وسال جا 


حاصل ہوگاء ا کی وکر جم یات انشاء الد تیا وف تا سا ینآ لی ر ہی ںگی- 


3 ور 


قال لابح الإ يدبن صمو لان حكمه ثبوت يد الاستیفاءء رالاسييفاء يلو الوَجَوبَء قال 
ا لۂ ريخل على هذا اللَفظ ان بايان القضمونة باتفا ن يصح الرهُن بها وَلَادَينَء ويمکن ان 
سارہ ان و وت جح درو ود۔ھ بر 3۔03 


يال إن المُوجب الأصلي فبها مو الْقيمَة ری سی یماح و 
تصح الْكفالة بھاء ون گان ا جب ال بعد لهك رلته جب عند لهك 27 السّابتقء وَلهٰدا 


و اوہہ ٹےو دورو 


يوم القبض فیکون رھنا نا بعد وجو سب وجوه قَيَصح كما في الکفالة لهذا لا تبطل الْحَوالة 
لاپ بخلاف لرَديعّة. 


رچه: وا می سکہ ومون کے بر نے شس ی نک ہوا E‏ وضصولیا یکا توت ہے اور استیفاء 
وجوب کے بعد ے» صاحب ہدابیفر مات ہی ںک ای لفظ پر ان اعیان سے اکال وارد ہو سے جو بز ات خو مون ہیں چنا چان کے 
و سے عا لان دی یں ےن ےک ہے جاب دیا جات ےکا اعیان ۲ل وپ س تست سے او رمیا کو 
وای کر چھککاراے اس اقصیل کے مطا بی یس با اکر ماع یں اور ست دن سے ای ییے ان اعیا نکا اد نے اور تمت 
اکر چ(شی مخصو بک )ہل رک کے بعدواجب ونی ےکن وہ پلاکت کے وق قب سال یکی وچ ےواجب ہو لی ہے اک 
مخصوب میس شض کے دو نکی تت مم ہوئی ے بداو ہ بپ وتوب NESE‏ موا جیا کالہ شش 
ہے اک وج ین مفو ب کے سیا تق تی رکرو حال ای کے ہلاگ ہو نے سے پاش لیس ہوگا برخلاف وولج کے 
اللات: 
وا ایا ہہ صو لکرنا۔ طیعلو بی بعد میں ہوتا ےل پآ جا ے۔ 

رک نون سے ومن کے بر نے می کا نے ۱ 

صور مت کل بی ےک امام قد ورک ول کی وضا حت کے مطا تی رم مون کک ہی رم نک ہوا ہے اس یی کر 
کم ہے کم نکو ایا فضعاصل ہو جا جس سے وی نکی وصولیا لیکن ہواور اہر ےک جصولیا لی ای 2 جب 
ا ے پیل درن خابت اور پت اورم کید ہوچاے کن صاحب باپ کوامام تد ورک وی کا رز اك نین ہے ای و 
فرمات ہیں کہ إل بدین مضمون کے زر لے جو ریا گیا ے وہ ناس بال ہے کوت وہ چ ہی جو ہزات خور مون ہو ہیں 
ےی خصو بک ا مون فی ذا ہوا سے اور ای کے یف س بھی 07 ہوتا ے عالاگلہ وہاں دان ہو معلوم ہو اک 
لايصح الرهن إل بدین مضمون کا حمردرس تکل ے_ 

ویمکن الخ آگے خودصاحب ہدارا یکاجواب دسیے و سے فمرماتے می ںکاعیا نکی بنیاد بے اکا لکنا ورس یں ے 


رر OER BTR i‏ یناو کرد RL‏ 
کیرک اعیان می موجب ای تمت ہی مو ہے اور جہا ں ہیں تی نکووائہ سکیا پاتا ےا وائہ لکرنے والا بر امہ ہواتا ے: 
:رمال اعیان مم بھی جب قبت بی صویپ ای ہے اور تمت دین ہو ے تو اعیا ن شوت کی دبین ہی کے میس رئ پا 
گیا ءادر جب اعیا نک کفال تچ مون ہے اور در نک بھی پیج مون ہے نے جس ط رح اعیا نرہ نک ہے ای طرع اعیا نک کنات 

بھی درست ےت 

ولشن کان الخ بیہاں سے ایک سوا مقد رکا جواب سے سوال ہے ےک مفصو بکی جس بھی اعیان می دای سے اور 
آپ نے قب تکومویچپ اص یق اردیکراسے دبن ایا سے عالاککہ ج ب کش مخصو ب پاق رہ ےکی اس وق تک ا یکو وا لی کرم 
رور ہوتا اورا لکی ہل اکت سے لے تم کو وجودجی یش رہتا۔ 

ا کا راب ہے س کیک ےی مخصو بک ہل اکت سے ممل ا لکی تمت گاکوئی وجو دیس ہوتا کین بلاکت کے بعد 
وپ یہت واجب و ےلو وان ال یک وچ ے واجب مون ہے اوران الل ی ایکا سج بکپڑاتا ہے فق کا ضالطہ 
ے ”المضمونات تملك بالضمان السابق “کہ بم شونا ت مان الق یک وج ےلوک اورمتبوش کے جات ہیں ء ای 
نیے بلاک شر وی مغصو بک جو تمت انی چا ے دہ وی تہت ہو سے جونحصب اور قضہ کے ون مو ے اپا اب شی 
مخصو ب راک عینش £ وہ اۓ سبپ ووب شی دن کے وجو کے گی اور ایام ړورک تی کا ی وک کہ 
الرهن لایصح إلا بدین مضمون اور طرش مقصوب کنا ہولی ہے اییے ا کا ںی درست اور چا ہوگا_ 

ولھذا الخ ا لکا ماگل ہہ س کہ جب ہے با تآپ کےد با می ںآ یک اعیا نہ شو یل اکل تمت ے اورمخصوب 
کی اعا نو میش وغل ہے و اس با تکڑکھی ہے ذا س چگ وک اگ رشی مخصوب کے سات حوال متیر ہو اورمخصوب 
لاک جاۓ تز حوال اٹ موک مشر مان نے سلرا نک یھی غص بک لی اورسلران کے ف ےی کا قرش ہے اورسلران نے 
اس قرش کی ادا یمان کے جوا ےکردیاادد یو ں کہا یمان نے یر یھی فص بکی ہے تم اسب قر ےئوس ا یکی یکو 
ان ے بصو لکرلوہ اب اگرنتمان کے پاش سے د ہی نا ببھی ہوانۓ نے بھی وال باشلا ہوگا او ری نمیا سے ا یکی 
تمت وو کر کات دارہوگا_ 

ای کے مرخلاف اگرنمان کت ال سلما نک یگھٹری ابات رکی ہو اود وہ پلاک ہوجائے چ رادا ن م سے بی کم 
نھان سے اپنا قرش سے لواو اب حوالہ درس ت یں ہے ؛کیونہاماخت ہلاگ مو ےکی دج سے وال پا و جا ا ےکی امامت یش 
وال امامت کے ساتھ ہے ن کال کے موحب ای لی ت کے ساتھ ہے۔ 


پ مص ر ودف ٹچ ٹا ےڈےسم سے ل e‏ 2ے اوو ی کاقاو ہے و و او ےئ 
فال وهو مُضمون بالاقلي من يمه وَمِنَ الین قاذ هلك في يد الْمرتَهنء وَقيْمَتة والب سَواء ار 
ڈودے وے واو رد نے ہے ےد و وو ور ےی یو ٹر ڈوو ےو ے۶ دوو 
المرتَهن مَسعوفيا لدَينه» وَان كانت فيم الرَهنِ أ كر قالفضل أ لان المضمون بقدر مايقع به الإستيفاء 

دورو و 5ر5 9و وسے ر ےو 


ہر سے ےد و ے دےےےد کی٤‏ يم ےہ ید ےو ہےر : ٌ کو کے 
ذلك بقدر الیْنء فان کانت اقل سَقط هن الذين بقدرہ ورجع ۱ تھن بالفضلء لان الاستیفاء بغدر 


4 ITT و‎ 


سس - 7ھ اہ ےہ 3 3 26 رر سے 
مله قال رر ری ْنَمو ية حتى لو مَك الرَهْن ريمت 


2 گے جلر(م) سا کچ رشن اورکروکی کے اجام وسال اگ 


الله > ٣‏ رظخےر۔ ا 


آلف رَجَع الرَامِنْ ن على الْمرتهنِ بس بان له عَدِ يٺ علي چ قال يردان القضلَ فی الرَّمْيء 


سس سی 


سے2 و ووو #@ پور ےووہ ر روہ 
اده عَلى الین مرهونة لگونها محبوسة مَضَمَْةِعَیبَارا بقَذرِ الین وَمَذهبتا مَرُوِىٌ 


کت 
٦‏ 
ج 
Cn‏ » 
a‏ 
۹ 


و 9 ر 


مرتهن يد الإستيقًاء ۽ لایو ج جب الصَمَانَ ال بالقدر 


1 
نيد ا 

الْمَسْتَوُلي ما في حَقيْقَة الاسْْقاء والزي ده مرهونة ضرورة اماع خيس الذَصل بدونهاء ولاضرورة 
فيحن الضمّان» وَالمَرَاد بالترادِ فِيْمَا رُریَ خَالَة ال ان روي عن انال المرتهن أمين فی الفل . 
رچه: فرماتے ہی کہ مرون رہ نکی تمت اور دن ہے اشن کے تیر مون ہوتا ے لزا جب مع رہون مرن کے م س 
ہلاگ ہوجاۓ اورا کی تمت اورد گی ن ای ہوں تو مرن اپے دی نکو وصول کر لے والا ہو چا ےگء او راگ رئ نکیا تمت زیادہ مونو 
زیا دق بات ہے یشون ای مقار ہوک تارمل اتنا وا ہواورودمقدارقرض کے بقرر ہے پچ راک رئ نکی ہت 
دیع ےکم ہو ای مقدار ٹیل دن سے ساقط ہوگا اور رہن (را ئن سے ) زیا وی کو وائیں ےک کیرک استیفاء مالبت کے ابت زر ہوتا 
ہے امام زفر ٹوا فرماتے ہی ںکہ رن مون پالقیمت وجا ےہ یبا لک کک گر کن ہلاک ہو جا اود ا کی تمت رین کے دن 
ندرہ(۵۰۰٥)‏ سو چواور و ین ایک نار وا راک ملین سے پا سووایں نے لےگاء ا نکی وم ل حضرتت نکی عدف سے وہفر ماتے 
ہی کہ را من اور م٤ن‏ ران یش یا یکو اک دوسرے سے وائیں یس کے اورا ی کد ن زياد ون ےوک زیا وی 
درن ک کون کول ہے ابدادہ دی نکی منقدار ےتا کے ہے شون ہی 

جماراغی ہب حطر تک راو ر حر کہ اٹہ مسحود نا سےمنقول ہے اور ای کیک مر کے وص ولا یکا ف ےء 
لپزا پوسو لکردہ مق رار س تی ا نآو واج بک ےگا ےق استیغا ء یل ہوتاے اور زیا ری رورت کت مر مون مون سے 

ھ7 س سے لخ لک ع ے اوران کک یی شکوئی ضرور تس ہے اور مام زوو کی روایت 09-1 لفظ تراد 
سے ئن کیا عالت راد ہےە ال لیک ترت کی تھی سے مردی ہے اھوں نے قرا اک مرن ذیادثی کے میں این ہے۔ 
اللغاث: 
رادان وای نادء ایک دوسر ےلووای ںکرنا- 

ارہ بلاک وچا ے و۴ تمت کات کے مواز دک پا نےگا؟ 

ال میس پودری شرع دسط کے ساتھھ ہے با تآ پ کے ساس ےآ پچگی ‏ ےکی ھرہون مرانک بح ہقبضہ ان ہوتا ے 
ھال سے اک کی مز یدوضاحح کرت مو سے فرماتے ہی ںکہ را نکی تمت اور ورہن بیس جن سک مت دارم موک شی مرہون اک مقرار 
کے ات شموں موک شلا اکر را نکی تہ پا ٭(۵۰۰) روپ اور قرش تن سو( ٣٠١‏ ) رو سی ےک مونو چ وکل دی نکی مقدارم ےا 
لیے مان اک مین سو )۳۰٣(‏ روپے کے بیقر ہوگاء چا ای رون مرن اګ ہلاگ ہوجاۓ اور ون اور د وولو ںکی 
تست برای ہوا معاءطرصاف رہ ےگاادررا جن اپ گھریرہ ےگا او من ا ےگ کوک صو رس ست ہبی مر نکا ا کوت ن ی چا ہے۔ 


ا سس لاو د بے ت ا پ 


ا و تھا ری ہما ےم i‏ 

را حتاف ی من کی کت ےچ وی انت ا ا 
جات گا اور را کوان سے زیا دی کے مطال کر ےکا ہن ہیں ہوا اس ل ےک اماتا ت میں ما نیل ہوتا اور پچ رھ ربکن بے اکن بی 
ار کون و ےنس سے وہاپٹا ن ن وہ صو کر کے لپا م رمو نکی بلا کت کے بع ر سط رب ران برک ال ذم موي 
اسی طرں مرن کی برک الم موگیا ۔ 

اورا رورت مال م وک رن نکی کون ےل ټډاوړر لز اده تک پوو ای ورت مون کے ہلاگ ٢ے‏ 
کے بحدراس مقت رارم دن سا وط ہوک تی مرہو نکی تج تھی اور با گی جود ہیں گا ا سے مرن داہن سے والں ےکا ای لی کہ 
استیغاء الت کے بتر ہوتا ہے اور یہاں چوک را نکی مالیت دبین سے نی اس لیے اسیا ء ےکا حق قن اورشیوت کے لیے مجن 
راگن سے زیاد تی کووصو لک ےگاء ٹیل وق رآ ہو ر احزاف کے ملک و نہب کے مطابق ے۔ 
امام زفر ا رکا لک اورا نکی رمل : ) 

ال کے پرخلاف ۱رت امام زفر ول کا لک ہے ےک رہ ںون پالقیمت ہوا ے او تیمت رن کے بق در ی مرن ب 
تیان واج وت ےی وج ےکہ لیم الک نکومرہو نکی تمت پنددہ (۱۵۰۰) سو روپ مواورق رش ایک جار (٭٭٭۱) مو یرم ر مون بلاک 
وجا ے نو راہن من سے ا ٭(۵۰۰) رو یصو ل کر ےک اور ہے جوز یادن موی اسے امام ت بج ےک رع لب یکوک یں جا ےگا۔ 

اس سللے میں امام زفر ویو کی یہی ول حر کی اھ کی حدبیث سے جومصنفعبدال رزاق میس مروئی س ےک یترادان 
الفضل یی را جن اور من دوٹوں ایک دوسرے سے ز باوث یکووالی ٹیس گے ءا کا ہوم ہے س ےک ارم کا د بن رک نکی تمت 
ےکر ات فا کن اون وان کےا کے او اک رف نکی مھ ا ران ےه رع کے وا لک کے اد 
یی یش دولوں برا بر ہیں۔ 

ان کی دمل مہ ےک ہیس طرح رمک نک مقدا مرن کے پام گہوں موی ہے ای طرح زیادٹی بھی ورین ےو وس 
مو ےاور چوک مق ھار را ٹون مون ےلپ از یاون ھی مون ہوگی او رع نون مرا کی وای لا زم اورضروری موی _ 

ومذھبنا الخ یہاں ے مار ر میا نیگئی ےک مکی ہے س کہ مارا جوملک سے وہ ترت کرای اور 
رت این ودنور سے مرو ہے اور ان حضرات کے ہاں کی رک کی زیادی کو امات می شا رکیا گیا سے چنا خی ت 
میں حضر تع راب کا یقول مروکی ے ”قال فی الرجل یرتھن الرهن فیضیع قال إن کان أقل مما فيه رڈ عليه تمام حقه 
ون کان اکٹر فھو أمیں“ ین 1گ راہ ن ا 02 بلاک ہوجاۓ اور وو رٹ ےم مونو مر نکو ا یک اورا دیا جا گا 7" 
زیادو ہو زاوی امامت سے شی اس لے میس مرن این ے۔ 

ووسر ی ی دل ہے س ےکم رمون پھر کی تہ وصولیالی ے اورقیض وصولیا ی کم ہے س ےک اک مق رار بی مو جب 
ان ہوتا سے جس مقدار یں استیفاء ہوتا ہے اد رتلا ہر ےک رہ نکی تمت کے زیادہ ہو ےکی صورت میس استینی کات زیر سے 
ٹنیس ہوگا اورز اد یکوامایت بی غا کیا جا ےگ اور گر بقول امام فر وی کے کم اس زاو کومرہون ما بھی لیس تو ا یک مرہون 
ہوا ی نیس سے بک ایک ضرورت کے گت ے اور وو ضحرورت ہے ےکہ جب دہ زاوی رون 209ء00 مون ےلو 22 


7 ادا جلر(م) ORI SOTE‏ کچ وروی کے احا وہای ٤‏ 
طرح مقدارد رن ھرہون ے اک ط رح بھی ھ رہ ون شار موی »یوک اس کے بخ رال من مق ار و نیگھبویں ی کیں موی اور چوک 
بیردرت عر ف “ی اور رک کے یں سے اس لیے ”الضر ورة تتقدر بقدرھا“ والے ضا کے قت رفک اور رک 
کے تی میں ا کا جوت ہوک او رطان کے یش ا کا جو یس وء یوک اس سے تخل لوی ضرور تی سے ٢زا‏ مقدار د نو 
صوحپ ممان موی نین ز یاون موجب ما نیش موی _ 

والمراد الخ امام زر وای نے خضرت کیاکی عد یٹ ے وا تر لا ل کیا تھا صاحپ بدا یہاں سے ال کی دی رر ے 
ہوم فرماتے ہی ںکہ بان عد ع شس تراد اور یترادا ن‌کا جولفظط اورم ے وہ مرہو نکو کے ےتا ےی اکرشی مرون 
کو روخ کیا ہا ےو ال صورت میس چوکی شی ہوکی اسے دائجن اورم نان ایک دوسرے سے وایکی لیس کے مان گرم رون بلاک 
بہو چا ئے لو اک م وی ے جو کم ے انگ سے اورا یکی س بی ےک دوس کی روایت میں خو رحط ےی زا 8 
سے میں م٤‏ ناوا ن قر ار دیا ہے اور راو یکی روایت جب ا کی روایت کے معارش ہو چھراس روای تکوتر ج وی انی ج 
کی کے مشابداورمتا مع مو کے ہیں اور یہاں ا کی دوسرکی روای تکو وک حطر تعراورحطرت این عو ی روایتوں ےم ر اور 
تقول ری سےاس لیے وی مت رہ گی۔ 


ت دروت 


قال وللمرتهن ان ب طالب الرَاهنَ بدينه و حبس به ن حف باق بعد الرّهيِوَالرَّهنْ َة الصَيَانة ق 


۶ اور ‌ َقَدّم. 


تمت َنِم به المُطالة والس جَرَاء الظلم قدا هر مطل عند لضي َحبسّة كما بسنا على التفصيل فيا تقد 
تنجد: فرمات ہی سک نکو کن ےکی دہ ران سےا لف رخ کا ہے تد .۔ ۱ 
ران کے بع ری مر کان با سے اور ئن تفا قد ت کی ز ری کے لے ہوتا سے اپا ای سے مطال یع ی بوک اورک کی سز | 
ہے بناجب تاصی کے پا راک یک کا الو لکنا وا ہک وشیا راکو ہرد ےگا اس تعمل کے ماق کے ہم ال مم 
ییا ن۸ گے ہیں۔ 
اللغاث: 
لاصيا نة پاش تک رناء ہیا [المطالبة پچ طل بکرناء تقاض کک رنا۔ مطل ال مطول _ 

زور ہے ہرود کل پ تفر : 

یق EE‏ ھک یکو پدکر نے کے لیے موتا سے ای 
عقر رن کے بح کی مر نکو میتی ماگل د جتا ‏ کہ دہ را جن سے اپ نے رت کا مطالہ ےکر ے او راگ ران“ نین 
کر ےن سید سے اگ فیا رک راد ے »کوک تر کی ادا گی میں بلاوجتا شجراورنال مٹو لک رن ےکی صورت یش مر نکی درخواست ر 
تی رام کوحوالا ت بی ڈال سا ہے اوراے ا یکا پوراا ار حاصل ے۔ 


372-٢‏ وڈ ہے 


واا لَب المُرتهن ديه یور ِاحْضَارِ الرّهْيِء ن قبض الرَّهْنِ قب إِسييقاء لايور أن یفص مال مَعَ 


5 ہے جلر(م) ی 


قیام يد الاسیْفَاءء ره نه یتگرر الاسِیْفَاءُ على اعبار لدل في د الْمُرتهن وه تا رادا احضره اهر 
هی سيم الذي أو ينعي حف گم تع حن هن تَحْفيْقً وة گا في سيم المي رامن 
تم يسَلَم المَن ارلا 
تر چه: اور جب مرن نے اپنے یکا مھا کیا و اسے رین کے حاض رک ےکا گم دیا جائۓ گا کیو قب را قیضہ 
وجصولیالی ہوتا ے برای استیفاء کے باق ر سے ہوئے مرن کے لیے اس مال پر فی ہکرت ہا ہیں سے کیہ (اییا ہونے سے ) 
وصولیا ی کرد ھو جا ےکی مرن کے کے میں پلا کک اتبا رک ے ہوۓ اور پاک تل ہے اور جب م٤ن‏ رک نکوحاض کرد ےو 
پیلے دائ کو رش سی دک ےکم دیا جا ےگا کہ مر ن کان ین ہوجاے چیہ کہ دائ نکا ن صن م وکیا ہے کہ با کی کا 
اللَات: 
إا ضار ما ض رک رن تا سماء پچ وصو لک ناء ا لکرنا۔ فسوی ہہ برا بک یک ناء با ہم ای ککرنا۔ 

دن کے مطا لیے کے بعد لے رہن تک جا ےگا : 

مورت ستل ہے س کہ جب هن داہن سے اہین تر کا مولا کر ے اور را ئن ارا ا رد خی 
.یی رن ےش مرہون کے لا نے اور ما رک مطالہ کے یرتک ی مرہون رمک کا تقب استیفاء ہے اور اس کے 
ٹیش میں مرو نکی پل اک کا اال کی ے اس لاگ احضارمرہون سے پیل مر نکوا کان سی فرش دید یا جات ےگا تو اس کے 
جن یں استیفا کرد ہوجا ۓگ اوران ییارگ راو رکیماٹ دونول مہ سے کروم ہو چاے گالپ ا استتیفاء کے جوانے سے را ئن اور 
من ٹیل مسماوات او تکر نے کے لیے پیل مرو نکوا حضارھ ہو نکم دی ات ےگا اور جب وو مہو لوحا رگرد ےگا تو اب 
راک کہا جات ےگا کہ بای ھت نکا قر ضہ اس کے جوا ےکر وو ہکیونگہ مرہون مو جوواو رشان سے اورتمہا ران ال ٹیش خابت سے 
امت کان اسے اس کے جوا ےکر کے اپناطق شی مرہہون نے لوہ یس با ع اورمشت ری می لبھی بی صورت مون ےک یل بل 
سے حاضرکر نے کا مطالہکیا جا تا ہے اوراس کے بع رشت ری سے پان دلوایا اتا ہے٠‏ اک طرع بیہا ںی احضا ر رہون کے 
بعد پیل راہن سے مرک نکاقرض دلایا جا ۓےگا۔ 


رد اھ رہ 


ے29 ر 


َاِنْ اله بالین في 2 المد الذي وََم عمد فيه إن ان الرَهْنْ معَالَاحَمُلله وَلموتة قدا الجَوَابُء 
اس تر و اد“ ر۸. 

لن امان كلها في سج سس ا" 

اء في في باب السَّلم بالإجُمًاع» ء وَإِنْ گان له حمل ومونة توفي دی َلَايَكلَفُ إِحْصَا 


او دو 9 بی مر 


ص683 ت 
هذا نقل وَالْوَاجبٔ عَليه الیم ب تی الخْلية رآ الل من تگان لی گان ضور یم 
ا 


ولم يرم 
ر چه: اوراگ رم تن نے اس شہ کے علاوہ س جہاں عقد وان ہوا تھا را من سے دی یکا مطال کیا تو اکر رک ان چزوں یش سے 
ہو کے لیے بوچ اورمشعقت نہ ہو میں م ہے »کوک جن چنزوں سل اورم و نیس ہیں ان می لیم ےن میں جملہ 
عقامات مقام دا حدکی ط رح ہیں٠‏ ی لے ہا ب الم یش ای چ میس مکان ادا اانا یں سے 

اوراگ رن کے ل وم مت موتو مرن ایتا رض وضو کر ےگا اورا سے رہن کے حا رکر ےکا مل یں بتایا ہا سے 
0 ہے عالائک من ی ی قل اجب ےک یک چک سے دوس ری چک کر ا ای سل کاک سے مرا نکو بہت 
زیاد ضر ہوگا اورال نے ضرر رواش تک ےکا لت رام می ںکیاے۔ 
اللات٘: ۱ 

حمل )!جه ڈمؤ ون شقتء ذمہ داری۔ الایغاء 4 ادا کی ایستو فی صو لکر کےگا۔ احضار 4 

ںکرناء حا ض کنا مود 

کت رفاسم ھت 
مطا ہکمر ے تو سب کے لہ ید یھا ہا ےکک رمو نکی در ےک چڑ ےن مارک گرم ہے اود اسے اٹھاے اور ے 
0 0/0 کر دوس ی شال ہوینی مرہون لی چ 
مل گی موتو تار ےکاسے نے جانے می سکوکی وشوا ر ی یں موی اس لیے اس سورت میں یہا ںجگی ویم ہوگا جوا ے 
پیل وا سے میس ییا نکیا گیا کہ پیل ٤ن‏ سے احضا رک کا مطالہ کیا جا ۓ گا اور پھر اسے اکا ٹر دیا جات ےگا یوی م 
کے جو انے سےتمام مقامات مقا م داع دی ط رع ہوتے ہیں ء برا جن ط ر متنا عق یس پیل مر نکومریہون حاض رک ناڑا ای طرں 
مقا م قد کے علادہ دوسرے مقا م می بھی ا سے پل مہو نکوحاض رکرنا ہوا اس کے بد ہی اسے ا کات دیا ا ۓگا یوون 
ان چرول کے کے مالاحمل له ولامؤنة ای لیے ان اشیاء س باب اکم کے اندرگھی متام ادا جن کی وضاحت ش نہیں 
ادتقا مق کےعلادودوسرئی بھی ادا شی موک ے۔ 

وإن کان الخ را 20 بھ "و" ھا ری کک رکم ہو اور اسے ایک چ سے دوسرکی چگ نے جانے 
میں ری اورمشفقت مولو ای سورت بس مک نکوا کا تن دلایا جا کا اور اے احشار مہو یکا ملف ہیں بای جا ےک 7ے 
اب مرون 6 احضارٹں برقل :و الاک مرن کے زرےصرف راہن اورممون کے ما شی ن ل کرنا واجپب ہے اور ایک چل ہے 
دور ےچ مر ہو نک لکنا واج گیل ہے ؛کیولکیہر ای میں مکی نکیا ضرر ےاوراں نے ضر رکا اتترا مکی ہے لیفرا مین سے 
رئ ضر کے بی ترا حضا رم یہون کے بخیربھی ا کان دلدایا ہا ےگا 


سر ڈو وس و ٠‏ 


وو سَلّط الرَهی ال على بيع الْمَرَمُون اة َد او َة جار لاطُلاقِ ار قَلوْطَالبَ الْمَرتَِنْ 


7 ا بل جک لب وا تھی یا اج رن اورگروئی کے احا م تال جا 
بالدين لایکلف المرتهن اِحَصَار الرهُنء نه فُذْرَةَلَهعَلَی الاخضار ۱ 
تر یل : اوراکر رام نی ماو لکوم ہو نکوفر شی برمسلطکردی اورا نے نظ ی اوحار یی تو انز ے یوک ام 
سے پچ راگ رم رہن نے دی کا مطالی کیا ا سے احضا ر رک کا مکل فکیل :نایا ہا ےک یوک احضاد پر ا یک فد رتنم سے۔ 
ا 3 
للغات: ) 
سط م اکا إنسیئة چ ارعار- 
رم نکی فرشگی: 

صورست ستل ےس ےک اردان اور ٹن نے انفاقی راۓ سے کی عاد ل ق کوم ہو نکی خر شی کا وکیل ب کرس کے و 
رتو کو رک دیا اور رائجزن نے ای س لوی مرکو کے کے کم دیدیا تو عاو لآ ر یکا اے نظ اور اوحار دولوں رح بنا درست 
0+ و سے لیا ای میں نر اور دھار دونوں طم کی فر شی شال ہوکی اورک جائز ہوگیء 
اب اگ مجن اس حال یش ران سے اس رکا مطال ہکرت ےا اسے ا ل کان دلا یا ہا گا اور ا سکوا حضار رہ کا مکل کیل 
7 میں کے یوک جب مرد عاو کو ای مر مہا اکر وا کیا ےا ظاہر ےکا بای مرون سے ا کی تد رت م موی ے اور ړو 
تہ رت احضاراوٗتلیم الکن ے۔ 
وگذا دا مر المرتھِنَ بيه اه ولم بض اَن نه صاز َي باع بام الراهن فَضَارَ گان اراهن 
رهه وهو دين ولو قبضه يكلف إحضارة لقيام البدل مَقَام المَبدل إلا ان الذي يتولى قبض الكمَنَ مُو 
?وو ٤‏ ر ر وو 9 ڈ5 9 و رر و وت سی و9 ای ےید وشو 
المرتهنء رلانه هو العاقد قترجع الْحقوق اليه كما يكلف إِخْضَار الرَهْنِ لاسِْيقَاءِ کل الذي يكلف 


م 


لاء جم قد حل وحمال اللاك تم إا ق الفمَنَ ومر إحُصاره اسيا الدیْيٍ لياه مَقَاَ 
2و 7 س, ہے بے رو ٹڈ وہ ٹ روودےے۔ ۶ر کو وو وو a‏ ار Ra‏ ےو 
العَیْنء ودا بخلاف مَا اذا تل رجُل الْعبْد المَرْهُوْنَ حَطا تی قضي بالْقیْمَة على عَاقليه في ثلث سِنينَ لم 
ڑے 7 ےت 56 7 9 ر روہ کس 3 ر ےو e‏ 9 وفے۔ ف 
جر الراهنْ لی قضّاع ال تی بحر كل الیم لن َة حلص عَنِ الرّهْي قَلابَمِنِْحْضَارِ كله 
کے قوج د و او وک ی ا ی ا و ت ج e‏ ا 
ما ابد مِنْإِحضَار كل عَيٍْ الرَن وَمَا صَارَث فة بفعله وَفِيمَا تفُم صَارَ كينا بفعُل الرًاهن قَإهَ إفترةًا. 
سصسممہجے م مہ ا مج ہہ و ا ا س ا ا _پ_ گے کک کے سے 
لز چه: اورا ہے ی جب ران نے مر نکرشن A‏ کن ن رش اء 
کیونکہدائن ےم سے یت ےکی وج سے مرہون د ہن وکیا اود ایا وکیا وا کہ ران نے اس حال یل اسے رہن درکھا کہ وہ در 
ھا اورا رین ےی ب ت ک رل تہ ا سے احضا رک۲ ماف بنایا جا ت ےک یوت برل سپ رال کے قا م متا موتا چمرک تین 
تعکر ےکا موی موک کیو وی عافد ے اپ زا ا یکی ط ر ف تقو ئن عار ہوں کے _ 


اورش سرع وداد بیع وضصو لک نے کے لیے مرک احضار رم نکا مکلف ہوگا ای ط رح اس ایک مکی وصوایالپی کے کی 
احضار ر نک مکلف ہوک یس کا وقتہ پوراجو کا ہو کوک ہلا کیت رہ کا اشمالی ہے چم جب مجن نے ین بے قیضہکرلیا تو د نکی 
جصولالی کے لیے اسے احضار نکا عم دیاجا ےکا مین ین کین کے قاسقا م ہے۔ 

از وک وات کے یتین نے عحبد مہو نکوطاً ات ا و ا ا 
ہق تکافیص کرد کیا ت راج نکوادائشگی دی پروی کیا جاک ٣‏ ص0 ری تمت حاض کرد ے کول 3 مت 
رک نکاہرل ہے لہندابیاری تست نو عاط رک نا رو رک ے کے ود سے رم یکو حا کنا ضرو ری ہےە+اور ہا ں تین رن کل 
ا یا سے اور ال سے پیل دالے مئل بیس را جن سیل سے رال د ین ہوا اء ا لیے دونوں کے ایک دوسرے 
ے دام و کے _ 
اللغاث: 

یتو لی پچ متولی ہوناء مہ دار بنا۔ إنجم چ قطاء حص 2 و۔ لإاحضار چ حاض کرناء ی یکر ناء اخ لانا_ الم 
یبر ورت لکیا جا ۓگا۔ 
ری نکافر ڈگ اسدی کا صیال:- 

ےچک اا ےک ہرد جا ف بپ اش دیک ووی مرہو نکوفروخت 
ےا ر کول کے اون بلتم میس مرہونکو چ ں کاس 5 تت بر فی کیا اور کرای سے اکے فرش 
طا کیا و اس سورت می بھی مر نکومرہون کے احضا رکا مکل کی بنایا جا ےگا اور ہروا احضار اسے اکا تن دیا جائے گاء 
کوک فک وچ ے م رمو کال را ردن وکیا ادر چوک اکا ہر ہونا رورا ےم سے ہوا ہےء اس لیے مالسا 
ہوگیاگوی کم ہو نک یکا دین تھا اور ران نے اک ححالت میس اسے رہن رکھد یا تھا اور ا ہرس ےک گرم رہون دن موت مطااب* د 
کے وقت ا کا احضا رض ور یی ہوتا اک طرح ورت ست مکی جب مرن رائمن سے ا دہ کا معطا کہ ےگا تو ا یکو 
احضارِ مہو نک ملف یں بنا جا ےگا ء ال اکر م٦ن‏ شرق مرہون a‏ وسو کرای موو ہپ ا ا و 
احشار مہو نکا 7 ءصءص-,- ‏ 0 ہے اور برل اور مد یکا گم ایک ہوتا ہے لپا ط رع اگمرمرہون 
موجودہوتا وا کا احضا رم ہن پرواجب ہو ا لیے ی مرمون کے برل بجی ن کا ا حضارگھی اس پر داجب سے بش کہ اس نے اس ہ 
بک رلیاہو_ 

ال أن الح ا تع یس کے وول تک رن ےکی صورت سے ہے سی اکر مرن ۴ و ن 
وصول نکیا ہوتو بعر یس استیفا ےک ن صرف اس یکو ہوگاء راا کڑس ہوگا یوک مجن ی مات او رمیا شر سے او رصقو کے مار 
ی کی طرف لو ہیں۔ 

وکما یکلف الخ اکا مال مہ ےک یھی تو را جن مان اا ار او رکشت وچا ے اور گی قط وار 
اک ا ہے فرماتے ہی کی ط رح مشت وال دین وصو لکمرے کے لیے بود ےم رمو نکو کی ین اس پور ےکن 


7 نال جلر(م) :1 کر ہر یھ یا کک دان اورکروئی سے کیام ومائل ( 
کو ما رک نا مرن پر ضروری ہے ای رح قط وار اوا وا یضورت کی تیا لرک ہونے بر لوقمت برای ا ۓآارے 
مرھد نکو مارک نالا زم ادرضرورک ہے ینک رہن کی ہلا ت کا اال ہے اور ظا ہر س ہکم رمو نکی پلاکت کے بح دران ایی 
ری ادا مکرنا از مکیں ہے چ جات ےکہ پپادی قط داجب ہو اس لے ران اورم تن می مماوات ثابت 9 اول 
کے طول کے وق تھی مان ب سے م رمو نکو حا ض رکا لازم اورضروری ے۔ 

وهذا بخلاف الخ صاحب غٹاہے ےکسا ےک صاحب پرانے نے وھدا سے او پر کے و کذا إذا أمر المرتهن الخ 
کی طرف اش روگ یا سے اراک عبارت سے اک و ےکم سے مین مرہو اروخ ت لردے اور پرا پچ 
قر کا مھا ل ہک ےا اکر رہن ےی ب قضہ نکیا مو ا سے انضارم رہون یا اضائیشن ب کدی سکیا ہا ےگا که راج احضار 
ھی رائکن پرااس کے قر شک اوا کی لازم موی کک ا قورت فش ین ن ورن کا بن زان کے ورای کک 
وچ سے ہے اس لیے احضاو رئ کے اخ رادا گی دی نکاخمیاز دا یکو نا ڑ ےکا 

لیکن اکر سورت مال وک لوی غلام تھا اور مرن کے الک ےط ا سے کرو پچ رقاضی تی کے ورثاء بے 
اس فلا مکی تمت واج بکردیا اور ای تیا کے اب سے تین سالوں می واک قب تک ملف نایا ا ب تن سما لعل ہونے اور 
فلام 1 ری قبت وصو لک ۓ سے یل اگمرم کین دا سے اپ نے دی ن کا ما ہکرت سے و نو راہ یکو ا یکی را کی واک پرجیورہیں کی 
جا کا ر م 07 e‏ تمت عاض رکا ےلو اک 
درن اسے ولوایا جا ےگا ور نیس کی وک ور رت مل ہبیش خلا مکی تمت اس کے کی کا برل ےہا رح استیفا ئۓ دہ کے 
یی پور ےھ کا احضا رضروریی ہے اک طرح می نکی ری قد کا احیضارجھی ضرو رک سے اور پھر نہ اس صورت میں مین کے 
و نے س را نکاکوئی ارہس ہے ال ےا انے ےکی ری تمت کے احضار ے یل اے دای دنہ 
کور کیا ہا اء اوراسی سے اس سے یس اور اک سے یکیل وا لے سے می فر بھی وکیا کہ پیل وا لے نے می ںین کے وین 


ix‏ س رام کا پا کے ےاور ہا یں ات 
ولو وضع الرّهْنَ على بد الْعَلِ ومر أن يووعَه َير قعل تم جَاء الْمرتهن يطلب ديه احضارً 
٤‏ سای سو وور مو وو .ار 


الرَهُنِ لان م وتن علي حيْتُ وَصّع على تد يره فلم ين تسمه في قُذریہ. 
ترنجد: 0 دی کے پاک دا رکھااوراے پم دی کک دوسرے کے پاک اسے ودلیعت رکد ے چنا نچ 
ای نے ایی ا کیا نچ من اپناد ن طل بک ےآ و اسے احضا رر کا مکل کیل بنایا جات ےگا یوک ای پر اخا وی کی گیا ای لیے 
ا اوران نے اس کے علاوہ کے پا رین رکا لپا دک کپ ردک تا یجن کے ہس می سکیس ر گیا ۔ 
اللغاث: 

ابو کہ 4 ا ںکوورلعت کےطور بر رکھواۓ 2 ومن برو یی کیا گیاء اتاو کی کیا E‏ 
کرتا سر دکرتا۔ 


)7 ا نْ اکا جلر(م) ES ED O‏ کچ رشن او کروی کے ا ام و سال چا 
رن دوسرکی جر لطور ایا جانے کی صورت : 

ستل ہے س ےک ای یتس ےکی سے رض لی اورت رض خواہ نے رک نکا مطل کیا کار دائن نے ای کے پا کی کک رسک سے 
انگارکردیا اور ال کے علاو کی آو یکو عاو کی ےکر اس کے پاک رشن رکھا اور اسے ہے اچا زت کی دے و کے ارتم موت سی 
دوسرے کے پاش مو نکولطو رابات رکھ کے ہواورائ تن نے ایا اکرگھی دیا نی مرہو کی یر ہے کے پاس رکم دیا کچھ راس 
کے بح رق رش خواہ نے را ئک اور دال سے ای رمک مطالہ کیا ت راان ج دای ہے اسے چا ہی ےک جپ چا پ حشرافت کے ساتھ 
ا کا رض اوا ء کرو ے اورا ے احشا ر رمک یک مکل ف شہ بنا ۓے و ا برا اتاد یکی اور 
ای کے علادہ دو سر ےآ وی کے پا کی دک کک تیر 8 کے پاس کیاد ی و ظاہر کا ےق رش خواہ سے احضا رک مطالہ 
کر ےکوی ن یں ے اور پچ معلا کے ت E‏ ےئگ جب قرش خواہ نے رئا اورمرہو نکیل ی 
ہیں وی آخ کے وہ اے حاضرکرےگا۔ 


سے ص مج رڈ َ5 پر وا سے بے رک صا و ا سا کا سی راوگ عدےے۔ 2 و 
ولو وَصَعَه لعل في يد مَنْ في عَیَالہ وَعَابَ وَطَلبَ المرتم تهن دين وَالَذي في يده يقول ودعي فلان 
راد ھا سہوے ہے سس ہو ر2 و 


دري لِمَنْ هو یُجْبَر اراهن على قَضَاء الین ن إحْصّار الرَهُنِ ليس غَلی الْمرَتَهنِء نه لم يقبض 
ناء وگذلك إا عاب لعل بالرَهْن وَلايدرى اين هر لما قَلتَا. 


ترزچه: : اوراکر مادقم نے ری نکوا ہیآ دی کے پاس رکھا جوا لک کغاات یس ہو اور عادل تا مب ہوگیا اور ٹن نے اپنے 
دی امیا یکی اورت کے پا رشن ہے دو یوں ہنا ےک فلاں نے اس م رے باک ود لیت ت رکھا ےاور یں معلو مک ہے 
رج ٰ000 ریو رکیا جا ۓ کا >کیوئگ رک نکوحاض رک نا من کے ذ ےکی ہے ای ل کاس ےکی چ زع 
فبضہ ی کیا اور ا ہے بی جب عادل رن نےکر اب وکیا اور ہے دلوم ہوک و ہکہال ہہ ال دک کی وی سے جم مان 
کہ کے ہیں۔ 
مرکو گے پرلفر: 

ہے وت ضف متا سک27 
و ادال کش نے ابی زی رفا سی تر کا معا کت E‏ رکھاتماوہ سن لگا کہ بھائی رہن فان نے 
ہیر سے پک ود اعت رکھا ےکن کے کش معلو مک وو سکا ےلو الک ورت بھی راہ اوش خوا وکا قرش اوا کر نے پہ 
جبورکیا جا ۓگ اور قرش خواہ ےک بھی نز کے احضا رکا مالک سکیا ہا ےگا ای س ہک صب ساب بیہا ںچھیا دہ بے باک سے 
اوران نے چ باک چڑ بض نیک کیا تو اسے حاض کیا خا کر ےگا؟ اور یھ یع اس وت ے جب مرو عادل رک نےگرفرار 
و ہے اورا کاکوئی نا ٹکانا معلوم نہ موتو کی قرش توا کے مطایے پرا ن سے ج را یکا رش اوا ءکرایا جا ےگا لماقلنا سے 
صاح بکتاب ے لأن إحضار الرھن الخ کی طرف اشار ہکیاے۔ 


ےد 


وا ا الذي أَودَعَة لعل جح الرَهُنَ وال ُو مالي لم َرُجع المرتهن على اراهن بِشَیٰء تی يت کو 
راء ته لگا جحد ققد وى الْمَال وَالتوٰی على المرتهن فَيتَحَقق إِسََيْفَاءُ الدين قَلايمْلِكَ لمال به. 
: وراک ووش رین سے اکا رکردے یں کے پا عادل نے رک یکو ولعت رکھا تھا اور وں کی کہ ی مرا ال سے 
۷ انت کن ا کان ک7 ےا اناد اوت اھ ا انال 
ہلاگ وکیا ادر ہل اکت مرن کے مون ہے ء ابا ترش کی وصولیا ی تق ہو جا ےکی اور مجن دن کے مطا لی ےکا زارکیں ہوگا_ 


اللَات: 


جحد اکا رکیا۔ اتی ) بلاک ۷وج استیفاء 4 وصولیا یا 

اران کر ہو پا ے کیا کیا جا ہے ؟ 

صورت متلہ ہے س کہ عاو لآ وی نے شلا فرب کے پا ما مہو کواما مت رکھا تھا کان فر بیدا سے کیا اور یکن لکا 
ک مر ے پائ لس یک یکوئی امام یں ہے اور جوکھی مال سے دوسب می را ذائی اوراپنا سے ذ ال صورت مس مال ہو نکوق رض خواہ 
کے امت بی ہلاگ مھا جات ےگا اور اسے را بن سے مطالبہ دک تن اک یں موک > کوک مو ورمع کے انار کے بعد ال مر مون 
ہلاگ ہہوگیا ے اور لاک کی قم دار ی قرش خواہ پر دی 02( سےا لی ےک رام رش وام کے ملاو تر ےآ ھی کے پاش جو 
رن وغیرہ رکا سے دہ ا کی او رق ر خوا کی ا تھا راۓ سے ہوا سے لپا مورت ستل یس شس طط رام ن کا مال ہل اک موھ ای 
ط رح رش خا وکا استیڈا بی م ہو جا ۓگ اور اے مطالب دی کاخ نیس ر ےگا ء ہا اگ رگواہوں اور وگووں ےق رش خواہ اس 
بال کا راک ہونا غاب تکردے اوروو لت کے پیل وکو محر وم اور کرد ےا اس صورت میس ا کان بای ےک یوت بال دن 
مخمون ہوح ہے۔ 

نوٹتٹ: 7 کرت کے خیوں مستلوں شون لکن رت ون اد شعاد ےء الاک وہ درتیاقت مرن بیس 
ے؛ لان سےا ی یل ھنم ن و مر رعادل ي 
لگ لرن في یم ليس علیہ ان يتا ِن الج حى ييه لن 3 حُکمَة الع الد 
الى أن می الین على ما بسا . 
تنجدہ :ہے ہی کار کک مرن کے تہ یش ہو بن پہ یےلا ذم کد ہ کہ وہ راا نکواسے ییک تد رت د ے بیہا کک 
کرای ا کا تر قد ادا ءکر و ے »کوک اوا کی دی ن تک رہ نوس دائ ما عم رکتا ہے :ا صمل کے مطابی سے ہم جیا نکر کے ہیں۔ 
را نکوفر وخ ت ںکیا ہا ےگا: 

بس طرع دا کن کے پاس مر ن کا مال کل دی کدی د ہتا ہے ای طرح مرن کے پاس راہ نکا مال کل را جوں 


رتا ہے اس لیے صا ف سیرک بات ےکہ جب دائن مرک نکا مال ےک فذ من رام نکا بال د ےگا ء ای لیے امام قد ورک وی 
را و و ر ادا ءکرنے سے پیش رمو لمران سے ےک ینا ادرف وخ تک نا چا ہے ات کردا 
جا ےگا »کیو ال اکر نا رن اور ای کے خظتداء کے فلاف ے۔ 


وَلَوْقَصَاه الیَْضّ قله أن حبس كل ارهن تی يَسَْوفِي اميا عار ر بحَبْس المع قدا قَضَاهُ الدیْنَ قل 
سم رهن لرن رال المع لہ یہ مس یہ 
پ سم و 9 


هن مَا فضا لَه صَارَمَستَوفیً عن اللاك بالقبض السٌّابق فان الثاني ! اسَتِْقَاء بعد اسيفاء قحب رده. 


تتجہ: اور اکر راہ نے مرک رن ادا کیا تو اسے ین ےک ماش یکووصو لک ےکک پور ے رہ کو ردک ےک کے 
قا لکرتے ہو ء پھر چب راک مر نکو داد ین ادا کرد ےآ مرن س کہا جات گا کید رن را من کے جوا ن ےگردو کیو مان 
من یمزال ہو چک ہے ا ھک اس کے خی کک ا ہب کلم سے بے ران اک وجا ےڈ ران مرن سے 
وی جز وائیں 72 جو اس نے مرک نکودیا تھا > کو لاکن تکی وچ _ےثبض ال ےم ا وصصو کر نے والا موی 
لإزادوماوضو لر احعتیذاء بعد الا ستیفاء ےا ی لیے ا کا وائی گرا صرورگی ب 
اللَات: 
فیحبس چ رکناء بن رکرنا۔ فی ستو فی 4 وصو لکرنا۔ ارال م مون کا اعدم ہونا۔ ا سج دالس لین _ 

ری نکی وا کی لج وراو ان واہیں اکنا رور ے: 

ورت ستل ہے س ےک اگ دا ئن نے مر نکواس کے قر کی دی وق یں دگیء بک ای یش سے چ دیا ذ مرن بر را نکو 
وای سکرنا ضرو رک یں ے» لہ ج بتک ا لکا پا راقرض وول نہ ہوجاۓ ا وقت تک امیس رہ یکا اوراخقیار سے کے 
مو رر ستل ہل پپورے دی نکی وصول یا ینک مرج نکوس رک کان ےہ الب جب دا من نک نکا داد من اک کے جوا لن ےکر درے 
مرن پلازم س ےک دہ بلا ہیں اک رک اس کے ہوا نےکردےە اس سل کہ ج چزرادائۓ را سے بای شی پرا قرضہ 
وسو کرت ورت ہوئی اس لےینتی ضار ”اذا زال المانع عاد الممنو ع“ ےنت م٤ن‏ رک یک پر دی داجب ے۔ 

فلو هلك الخ ا کا عاص٥ل‏ ی س ےک را٦‏ نے فو مرک قر اوا کروی کن مر نکی جاغب سے سیر وی را سے یل 
ھی ران بلاک ہ گیا ے اب دا نکو یقن ےکددہ مم نکودیا ہوا یال وایکی نے سے »کیک رک کے بلاک ہو ےکی وج ےھنن 
بی اپنا تن وصصو لک چا ےء اس لیے ا ب اکر دو ایتا تن وای یں کرتا تو یڈیل وسو لکرن وک اور ایک کا ومحوش ہونا ا زم 
آ ےلاو ارت ےکن سے اس لورت مستلہیش مرک برا ن کان وا ںکرنا لازم ے۔ 


و ذلك لو تفَاسخا الرَهْنَ ل حَيْسْهمَالم یقبض الدينَ أو ر سر يبطلا الرهن إلا بالرد على الرٗاهن على 
د 


۲ 


وجه الَْسخء .له قى مضموت ماقي ابض وَالڈينْء ولو عَلَكَ في تد ده سقط الدَيْنْ إا گان وَقَاء بالدين 


لم ادا جلر(م) 7 XS‏ سج اک ران او کروی کے ا ام سال جا 
لاء الرهن. ٠‏ ۱ 
تسچ : اوراے ہی اکر راجن اومن نے رھک کیا ت مہ نگل را ہکن مکل ےہاک ےکر دہ دن ےر 
کر نے یادا لوا ی سے بر یکرو ے اور ران پا لیس ہوا ران باطو واچ ںکر نے کےساجہ اس ل ےک ج بتک فی 
اور قرش بائی د ہتاے اس وفت کک رہ کی مون با رتا ے اور اکر رہن مرن کے قبضہ یس بلاک ہو ہا ےت رض ساقط 
ہو جا کا یش شی ران با ہواوراس سے دی نکی ادا مگ یکن ہو۔ 
عقر رک رخ is‏ ورت TATE.‏ مر ے: 

مورت متلہ ہے س چک اگ راہن اور مرن نے اھان دائے سے ذبا طود رئ کور کرد یکن راان نے مر کا دن 
وا نی کیا اور تی مجن نے را نکود بن سے بر ی کیا تو کی کی ا ےکی رک کان حاصل د کاود ج بتک رک برع جن 
ضر ہک سے یا را کو اس سے برک کرد ے اس وق تکک ا لکا یقن باق اود برر ار ر ےکا باو ان و نے 
عقر رئ اع ل یں ہوگاء إا 6ص ۹۹) 
ج بتک رن پمک نکا تت برقرارر گا اور درن پر راہ کا ہر ےگا اس وش ت کک رہ کی مون ر ےگا بی وج ےک اکر 
انس مال میس مین کے فقیضہ میس رن ہلاک ہو جائۓ اور رن اور و نکی لیت برای مولو دجن ساقط ہو ہا ےگا یوت رن با سے 
اور درن ا یکا مقائل ہے انارک نکی ہل اکت دی نکی ہل اکت شا ہوگی اور راک برک ال مہو چا ےگا 


لیس للمرتهنِ ان ينتفع بالرّمْن لَاباسْيِخدام وَلاسُکلی ولا لیس ا ان يَأَدَنَ لَه الماك لن ا 


الْحَْسَ دُوْنَ الإنيقًاع» » ولیس .ا زع یوون وای رن لال کر تی1 
ي. 


ر ر 


ولاية الإنتفا ع بتفيه فَلايَمِلكَ تَسْلیٔط غَیْرہ عَليهء قن فَعَل گان معدي رأايبطل عَقد الرّمْن بالَعَد 
زچه: اور رہن کے لیے رن سے اشا ےکا ح یں سے ضا خدمت لین کے طور ےہ راش کے طور براورنہ سے کے طور 
بالا یرک ماک اسے اجازت دید ےکرک مرگ صر ف س کان ہے نہک اشفحا کا ءاوررائی نکی جانب سے مسلط سے بخی رمک نکو 
ران کے کا کی نیس ے اور نی اسے اجادہ اور عاریت پے دیے کا جن ہے یوک جب اسے مات خود اتا کی ولا بہت 
نیس ےا وہ دوسر ےکواس پر مسا اکر ےکا کی با کک یں ہے او راک اس نے ای اکیاتذدہ ز یاو ی کر نے والا ہوگا اور اس تعر یکی 
وچ سے عقر رین اع لکل ہوگا_ 
اللغَات: 

طاینتفع بچہ فدہ اٹھاے۔ استخدام پچ خدمت حا لکرنا۔ اس کی )ہہ رش رت ننا 


لیو اجر کراپ دیا یر )اریت پردینا ظامتعدی تاوز_ 


3 اکا جلررم) OX‏ ہہ س۱ کی اک Sn‏ ایام ال چا 
ران ے فا مدواٹھانا درس تگڑل: 

سے شس ات ی و ا 07 
سے چنا ارہ لام ہو مجن کے لیے اس سے ضرمت لی کال نیس ہے او راگ رہ نگ رہ وذ اس می پان کان یں سے اور 
اگرمرمو نکپراہو تھا سے بین اوراستعا ل کر ےکا گنیس ہے ءکیونکشی مرہون میں مر ناوصر بی کان ہے ا فا انیس اور 
اس دام ویرہ امل اتفاع ہیں اس لیے یبس ب موم ہیں۔ 

ولیس له ان يبيع الخ فرماتے ہی ںکہرائ نکی طرف سے اچازت او رسلا کے شی رت نے مان رک عکوفر وخ تکرک ے 
تراک اسے اجارے پد ےک ہے اودتہاے عاریمت برد ےک ےکرک جب ازخودھ رج نکو رہن سے اتا عکا الان ۓے 
و پچھراے یق کو ںکر ہکا ےگوہ ووسر ےلوا یکی اجازت دےء تا ہم اگ یجن ای اکرتا ےو پاک موی او 
وزیادثی ہےمنین بج تھی اس کےا نل سے عق ر٢‏ نکی کت کول ایس ہوگا اورعقدجو لکا تس ہا رےگا۔ 


ر 2وو اط 


قال وللمرتهنِ أن بَ حط اله تم وروج ووه واوو الي في عَټالهء قال اه مناه أن يون 
ولد في عَيلہ ياء رَهدًا َي اانه في تدم ضار اديه وان ڪڪ بعر من في يال ار اودع 
صن وهل يضمن الثاني فهر على الخحلاف وقد بنا جَمِيْعَ ذلك بد ليله في الَرَديعَة. 
تنجد: فرماتے می کن کے لیے جا س کہ وہب اس خود رئ نکی ناش یکر ے اور ای یوک سےکراۓ ء اپل کے سے 
گراے اوراۓ اس نخادم س ےک رائے جوا ںک یہت میں ہو صاحپ ہدایفر ماتے ہیں ا ںکا مطلب بی ےک کا کی ا فا ریت 
یش ہوء اور م اس وجرے ےکن راک من کے فض یں ابات ےء پا ود یی کی رح ہوگیاءاوراگ کی ای ےآری نے 
رئ نکی طفاط تکی جوم تن کے عا ل ٹس نہ ہو یامن نے رک نکوودعت رک دک تذ و مضا مرکا او کی دوس بھی ضا نہوگ تو 
۱ کف فیہ ہے او ام نے ان س بکودائل کے سام ود اعت مین یا نگ/دیاے- 
رک نکی ناق ت کا یحم سکوحاصل ے: 
صوریب مست لہ پاک وار اور سا نا ےن مرکا نکی ٤‏ سی َو 

سے تاق کے اپ زیر میت اپ لک اور نادم سے ا لکی اض تکراے اد بن اسے فیا سے بے ر کے یوت 

کل د مرن کے قضے س امامت سے لپا جن طرںح وکر امانا تکی تفاظت ومیا شت ضروری ہے اىی ط ررح ا لک بھی جفاظت 
eT‏ ا ےش کور نکی کے بعال برمقررکیا جواس کے عیال ںای تھایام رن ن کک کے 
ال اس ود بجت رکھا اور کرای نے رٹ۲ نکوضا لع الا کروی تو ای کے سے دارک مان ب عاد ہوگی اورم رون تی مجر شا کیا ہا سے 
ک اراک پرا کا ضمان لازم موک کن اس کے اتات دوسرے پریکھی مان واجب ہوگا انیس ؟ تو مت لخطلف فیہ ے چنا اام 
اض وی ے یہاں ددسرے بان یں واجب ہوگا ج بک حط رات صا بن ک2 یہاں دوسرے کی نان واجب ہوگا ءصاپ 


ایی فر سے ہی ںکہ اس مک ےکی پو ری وضاح کناب الود جت یل ت )کر کے ہیں +آ پ رور اضرو ر ا یکا مال غر ا ۔ 
لوٹ: وا ر کہ ہا فی عیالہ سے مراد ہے س ےک کا اور فلا م مرن کے ات ر اش پڑ ہو ں خاو مرن برا کا فق ہو ا دہ ہو 
اس ےول بج کل ے۔ 


وَلأمَانَاتٌ تَضمنْ بالتَعَدی. 
:او جب مرن نے ران میں تعر کی مرن تا قص بکی ط رح ا نکی پورکی قب کا ضا ہوگا کیو مق راد ین بے 
جوز یاد سے امامت ے او تد یکی وجرے ابات بھی مون ہو یں ۔ 
علا نک کوتابھی سے رک جلاک موگیا: 

ستل ہے س ےک اکر رہ یس مر نکی طرف ےترک اورز یرل RI‏ شس طط رخ غص بکردہ چڑی یری تمت اب 
پرواجب مو ےا ی طرں عرین ب پپورے رک کی کی تمت واجب موی وئ ار چ قار را پ جوز ونی ےد ابات سے 
اور مان یکا صتا یی موتا رسو رت ستل میں وہ مو نکی طرف سے تح رک بای ے اور تحر یکی صورت یسا مان کی شون 
ہولی میں اس تخر یکی وچ سے ان پہ لور سے رک نکاعتمان و اجب ہوگا۔ 


ا سے کت 


و سر ےی 5 ٹے ‏ بور 2ے 8 ورس د دے کی مدع 727 درو ہے گر ا 

الو رف اها نمی في رة فهر امن ته ميجر با اع مال نه عير ماڈوں یو و اتا ادن 

قب و کو سء رھ کچ کے د و ا ا رجہ ےر سو 

بالحفظء والیمنی والیسری في ذلك سُواءء لان العادة فيه مختلفةء ولو جَعله في بقية الاضابع كان رھنا 
کی س وٹر و ENI ENC TS‏ 


مس .ھ5 گذلك تما فک“ 3ص 4 پا سر رد 8 سے ے3 
بما فيهء لان لايلبس كذلك عَادة ن من باب الحفظء وذ١١‏ لطٰيلَسَان إن لبِسَة لیسا معقادا ضمنء وان 


رَه لى ابق لم يضمن 
ترچه: پک رار ران نے مرون کے پاس اوی رک ری اور مجن نے اسے ای خنصرمیں ڈال لیا تز وہ ضا ہوگا ءکیوکنہ 
اتا لک کے ووز یاد یکر نے دالا سے ای ل ےکا سے استعا ل کر ےکی اچاز ت یں ہے اجاز تآ صرف حا ق تکی سے اورال 
سال یں دایال اور پایاں اھ برابر ہے کیو انی نے میس لوگوں کی عاد ت لف ونی ے اور اکر اس نے دی رانگڑیوں میں سے 
ڈالا تو وہ اک مقدار کے سساتج رن ہوگا جس میں ہے »یوگ عاونا اس طر اوی نیس یی جائ ےب تفاظت کے باب سے ہوگاء اور 
ا ہے بی اگ رمق وطر لے کے مطا لق جیا در یی ذ ضا کن ہوگاءاوراگمراسےکنر سے ب رکا تو ضا نیس ہوگا۔ 

ا کی ۔ جنر 4 گی ئی یں تہ ۔ وریہ با یں اھ ۔ اسان پچ رر ھی اد 


7 آنْا ہل جلرڑم) 4 7ر ےم اتب یب 07 کک ران اورکروکی کے اکم دمسائل جا 
کی اور چا در کے رہ نکا استعال: ِ 

بی بات آپ کے سان ےآ یی کردا نکی اجازت کے یرم تون کے لیے مر مو نعکواستھا لک نے اوراس کس یبھی 
طر کا تر فک رک اغتیا رڈ ےہ بی دج ےک ار را من ےکوئی اوی رن رھ یھی اور نون نے ما وط ر ہے کے مطا بی 
ا سےا ئی خض ریس بای نلیا تو وہ ا کا ضا ن ہہوگا یوت انس نے ہو کو استما کر کے اس میں نر یکروک ے اور ا ے تعر یکا 
یں ے اوراستما لک بھی اجاز ت کیل ہے ء اس لیے اس رال واجب ہوگا- ۱ 

والیمنی الخ فرماتے ہی کم رہن خواہ دا ہیں پات کی خص میس اس اگ یکو بین یا ایس تھ کی خص میس دوٹوں صورتڑں 
بش اس برعمان واجب ہوگا یوت رخص میں انی پہننا خاو سے اور بین وکو ںکی عادت ےک کوک دای بات ھکی خم میس تا ے 
کوئی با یں پات کی ای لیے وجوب مان کے لیے دا یں با یں سکوگی فر ن یں ہے ہاں متا وط ر لے پا سک یہنا شرو سے می 
وج ےک اکر من نے خنص کے ملاوہ وکر اگیوں میس ےکی الگی میس پپہنا و چک ہے ینتا محا یں سے اس لیے اس صورت میں 
اس برا نکیل واجب ہوگاء کے ہو د 

وکذا الطیلسان الخ فرباتے ہی ںک۔اگ ری نے متقادطر ہے کے مطابقی را نکی پاد رکو ین اوڑ لیا تو اس برمان ہوک 
اوراگر خی رمق وط ہے بے لن یکند سے پر ڈ ال لیا و ا نکش وک کوت خی رمتا وط رٹ مہو نکا استعال وجب مھا نکی ے_ 
وأو رَه سيقن أو اة دحا لم يَسْمَنْ في الاک وَضَینَ في ايفين ن اده رٹ بین الشجُعان 
تیجہ: اور اکر ران نے دو با نوا رگن رکی اور تن ا کے یں لکا لیا تو تی کی تصورت یں وہ ضا یں ہوگاء 
الہ وولو ارو ں کی صورت ل ضا کل ہوا > وگ وراي جک رووا رلک بیادروںکی يارت ہے او رین وا ری ا نے 

مإسیفین چ ولوار یں تقد کک :لوار ما لکرنا_ 

دوکی ہے نلوا ری لڑکا نا ترک ے: 

فرماتے ہی ںک اگ ردان ے گی کے پا دو با خی نگوارطوررن کی اور من نے ان یس نر کروی و بد یکھا جائۓے 
کک دہ تصرف مس در ےکا ے ار اس نے دونوارمیں لڑکا میں تو اس ےمان لا زم موک >کیوک دونکوارلڑکانا مقاد ہے اور جک میں 
پہادرلوک دونکوار اکر ما بلہکر تے ہیں اور گر اس نے ین وار یں لڑکا میں تو اس پرعضماننجیس موک ہک وف ین و ارو ںکولڑکا ےکی 
عاد تال سے ناو رم یل اور نکی زم کل ۔ 


2+ 2 ا کہ مرج 


۳ 7 وب تہے۔ ۶ہ ا 2 سے“ س پا گر رھ لے راد ےی ہے رر کڈ 5 
وان لس خاتما فوق خاتم إن كَانَ هو ممن یَتَجَمَل بلبس خَاتمینِ ضمن, وان كان لایتجمل بذلك فهو 


حافظ کک 
رچه: اورا مرن نے اوی اوی یہی تو اکر وہ ان لوگوں میس ے ہو جو وواکواھیاں ا نکر زیمت انتا رکرتا ےلو ضا 
ہوگا او راگرالن لوگوں میں ے ہو جوا ی سے ز ٹیس افیا رکا او ضا نیش ہوگا۔ 
وحمل چ ینت حاص لکرن, نواصورت مناا- 
اگروواگوٹیو ںکی عاوت ہو: : 
7<7ھ7ھ ےکن زی ےی جو و کے ےکنا ہواورای نے ایک ای 


پل ےن ری ہو رن نکی ای بے پر ضا کی کین اکر وو دای ےکا عادی ہرس کے نواعت شور 
کیا ہا ےگا ءاور ای برا نیل موک _ 


لاد 98 درد و 7 7 و DT‏ و قب ا 2 ر ,د 
ال وَمجرَةُ اليب الذي يُحْقَظ فيه ارهن عَلی المرتهن ركذلك أَجْرَة الْعافظ واجرة الراعي وَتَقَقَة الرَهُيٍ 
علی اراهن رصل أن خا ر لیل لري ر یه ُو على الرَاهن سَرَاءُ گان في الرّهْنٍ قضل 
0-207 دے 9 ے مجح ر یئ وو 


ا خلا الین باق ٤‏ ی ملکه و ذلك مَتافعة مه FE‏ یکن اصلاحة وتبقیتة عليه لما انه مونَة 
و و و مو 


روو ہی 


ملكا ا ف ر کر ا اه عَلْف الْحَيرّان. 
تر چه: فا ے ہی کا کرک ارت جس میں رن نکی تال ت کی جا گی مرن بے ہوگی اور اہیے ت ی گرا ںکی اجر بھی 
(ای بوک )ادر چوا ےکی ارت اورک کا نفتہررا “ن پہ ہوگاءاورضائیلہ ہے ےکرک نکی اصلاںح اورا یکی ابقاء کے لے نس چ 
کی ضردرت ہوا لکی ابجرت ران پر ہوگی خواہ رہن مین چ یادن ٢و‏ یا توء ای سل کین ران راج نکی کیت پر با ر ہنا ہے 
اور ای کے مناخ ای موک ہو تے ہیں لپا ا یکی اصلا کر اور ا کو پاق رکھنا کی ای کے ذے موک ہکوہ وہ ای کی ملک 
کی م مت ے جیما کہ ود اعت میں ہوتا ے اور پال کات اورپۓے می نفک طربح ے» اور دا ےکی اھت ای ن 
یش ہے اس لی ہکوہ بوا نک جار ے۔ 
الات : [ 

راع ی کہ چوا 233 وہ دای وم درک ما کل پکھا نا خوراک۔ فَعَلفٔ الحیوان پ4 
چانورکا چارہ- 
ا ور 

مورت سل ہے س ےک دہز یں حن مرہو نکی حفاظت سے ہوگا ا کا نان وق مجن پر اجب ہوک یوی ناق ت کی 


9 اپا AGRE SSE:‏ رشن اد رکردیی کےا ام د ئل جا 


تا و ے دار ی مر نکی ہے اسی ےک مس رہ نکی تفاظ کی جات گی اک کرای ہاور جآ وی رک نکی حفاظت اورک ر انی 


پ4 ماسورکیا جا ےگا ا کی اججرت م٤ن‏ کے ف سے موک ءکیوکہ ہے دونو ںکام ازكیلِ نتا میں اورتفاظت مرک کا کا م ے لزا حاظت + 


کے جوانے سے چی ںآ نے دالا رف چاورص ذ مجن کےسرہہوگا۔ 

اس کے مرخلاف ہردہ چ زک احق م مو نکی اصلاح اور بقاء ے ہوگا ا لکاصرفراورخر چ را کین کے ڈے ہوک ای لیے 
جوا ےکی جرت اور رئ کا فق راہن کے سے کیو ین رن رام نکی لیت پر باق د ہنا ے اور رہن کے مداع بھی راان 
ےک لول ہوتے ال اوررل یکا فق بار وه جاور وڈ ال کے وا ےکا نفقہ چوک راہ نکی کلیت ن رن یک مو ہے کیل 
سے و تے میں ءال لیے ا نکا خر چ گی ران بی برداش کر ےگاءصاح ب تاب والأصل ان مایحتاج کے ذر بی ہقاعدہکل یکی 
کل می ای مس ےکو یا نکیا ہے سے رام اروف نے دضاحت کے سات ر آپ کے سات یٹ کروی صاحپ پرایے نے کما فی 
الوديعة ک کر ا یک یکی چ کر ری س ےک ط ررح ودیعت یس اتیل نظ ا شا ءکا لفق رپ وتا ے اور اصلا ‏ دبقاء 
وال چڑوںک افق وور ء ہوتا سے ای طرں رمن یں کی جنا شت وا ی چو لکا صرف مرن بر ہوگا او زاصلاع وبقاء وا ی ایا کا فق 
ران ہہوگاء اور بیقر الیما ےلیم اک ری کےکھانے اور یی ےکا نفقہرا ن کے ز سے ہے ایی بھی چوا ےک ا فقراورای کی اترت 
بھی 9۳ د 1 0 


ومن هدا الجنس كسوة ایق وار ظثر ولد الرَهُنٍ وسقي مسان وگری الم 0 خی 
وَجُذَ وَالقیام بمْصًالجه.. 
تنجد: اوراس ی٢س‏ سے غلامک ہے م رہوان کے پچ کے لیے مرضع ہک ارت ہے با کی جال ےہ ر یکعداکی ے٠‏ 
با ے در خو ںی 2 ہے ا ںکا کک لاوراک کے دنک مما اجام دینا ہے۔ ۱ 
اللاٹ: 
رھبا ری لپچ رو ں کنا ورال و 
پیرکاری - داد شل ل 
لت 
من هذا الخ ٹیس اکا مشا رالی اصلاں او ریت ے او رپار تکا A‏ و 22 
دا ےکی اجرت م رہون اکر پار ہوا ا کی سی ی کی اجرت اور 202 کی ضرورت وتو ا کا صرفہ ای طرح 
تار درخ تکا صرق چا ڑن ےکا خقرادران کے علادہ 0 صرفج نک اتان مہو نکی اصلاں یہی سے برا مر 
ران کے ڈے ہوگا۔ 
فا ےکی ہی کور کے مادودرضتوں بن رکاش وف ڈالتا۔ 


7 


وکل مَاكَانَ لحفظم أو لڈم إلى يد المرتهن او رڈ جز منه فهر عَلَی المَرَتهنِ مدل أجْرَةِ الحَافظ ان 
ےہ rG Ye‏ َ‫ د مآ د ا ےی ےا ہے ںے لد 78 کد شً, 23 وو۔۶ یھ 9 
الماك حى له رَالحفظ راجب علیہ فيكون بَدَلَه عَليہء ركذلك اجره ليت الذي محفظ الرَهَن فيه 
وها في اهر الزوايةء وعنةأبي بوس وما أ راء اى على اراهن رة النفقة أنه سعی في 
تبیه ومن ها افم جعْل الاب فاه لی المرتھن نک مُتَائج إلى اة َد اوسْييمَاء اليي گان له 
رده قكاتت من مُونَة الر3 رمه وَهٰذا اذا كانت قيمة الرهن والذين سَوَاءٔ 
برنجد: اور ہرد ہکا م جوم رہو نکی نات کے لیے ہو با ا سے مرن کے پاک وائی کر نے کے لیے ھ یا مرمون 29 
وا کر نے کے لیے موود مرن کے ذ سے سے تی ےک را ں کی ارت کیرک اس اک مرن کان سے او رھاظ تکرنا ال ےو اجب ے 
اط کا عو بھی ای پر موک اورایے ایک رکی اج بھی مین پہ ہے جس میں مرم نکی اق تک جات ہے اور اہ رالروای 
کے ممطا بی کے 

امام ابو لوست لٹ سے مر وک ےکہمکا نکاکراریداہن پر موک افق کے در ہے بی ں > یرتک یع ہو کو ای رک کی سی ے۔ 

اورا یکم ےآ ب کاک لبھی سے چنا ہد رہن داجب 020ھ استیناء کے اعا ےکا ضرورت مد 
ہے جواسے لے حاصل تھا ء کہ دہ رمو کو وای یکر کے لپا یے ردکی مت میس سے ہوگا اس لیے ھرقون برلا ذم ہوگاءاور یگ اس 
صورت مل ے جب ر کن ادددی نکی تمت برابرہو- 
اللغاث: 

لإ کراء المأوی پچ مکان وک نکاکراب۔ اسي ار سکرنا۔ تبقیة ہہ باتی رکمنا۔ ا حعل البق وڈ ے غلام 

کووائی لا ےکا الام وھ نة 4 مشقتت»ذ مدای _ 
رم نکی حا قت کے ہے اورامام ابو لوس فکااخلا ف: 

ال سے پیل دضاحت کے اتک یہ با تآججگی س کہ ہرد ہکا م جومرہو نکی حطاظت ےتا ہوا کا خر چ ہاور صرق ہاور 
ا کا مکی اضجام دی من کے ذ سے اجب سے یی وج ےک ہاگ رم رون چھاگ ہا سے یا ا یک کوک جز دع رد ہوجاۓ اور اے 
من کے پا کی لانے میس یھ وصرف ہے نے دوص رذ ہین کے ذ سے موک یوک مر مون ک ےگس اور اس اک کا عق مرٹن ب یکو ی سل 
ہے اورا یحو سکی وجہ سے اک پر رک نکی طفاظت واجب ہے ءاہراعفاظت کے جوانے سے یی ںآ نے وا ےتا ممصا ف کی ای ےر 
داجب ہوں گے ای لیے خلا ہرالروا میس اا یک کی اجر تکوگھی ٹن ہی یہ لاز کیا گیا ہے جس می مرہو نکی حفال تک جاتے 
گی کوک کی من باب الحفظ سے۔ 

وعن ابی یوسف شر الخ را مہ نک طا ہر الرواے س نر مان حذ کا کراے م٤ن‏ بواج بپکیا گیا ہے مین وادر 
میں امام اورسف ولچ سے قول ےک مرکا ن فاش تک کرای ےرا ن پر واجب ہوگاءکیونک جح سکی ط رح قر سے مرہو نکی اصلاح 


7 ناب جلر(٣) SIOR‏ اک یک رشن اورکردئی کے احم وسا بج 
اورحبقی ت ”قصوو ہے ای طط رع مکان ےکی ال لکی اصلاح اورحیقیت مفقصود ے اورفقہ چوک راجن پر داجب سے اس لیے مکا کا 
کرای کی ای کے ڈے ہہوگا۔ 

ومن ہذا الخ ا ل کا اکل ہے س ےکم رہون غلام ہو اور وہ ھاگ جا کے نو ا سے وای لا نے ےکی ا جرت اور زددرگی جو ہوئی 
سے اس فقتہاس ۓکرا مکی اصطلاع میں ہت کہا جانا سے اور یٹیل ہشن بر واجب ے کبوکہ بچھاگے ہو سے عبر رمو لواپ لان 
باب تفاظت یل سے ہے اور مرک نکو ا یکی عاجد ت بھی ہے کہ جب فلام وای آجاۓ تو اکا چیہ والا قبس استیا ء شا بت 
ہوجاۓ اود ران کے مطالبہ پر وہ اپنا تق ےکر غلا مکو وای یکر کےء اس لے ”تع“ رد کے مونت می ا کیا جات ےگا اور چوک 
رد کے ت۷ م ضار ف مرن کے ذ سے ہیں٠‏ ال لیے صر کی ای کے ذے ہوگا۔ 

وہذا الخ صاحپ پرایفرماتے ہی ںک مرن پش کا ےو جوب اس صورت ٹل سے جب د بین اور رک نکی ست برابر ہواور 
اگکررگ نکی قبت و نکی تمت ے زیا دہ ہو کیا ہوگا؟ کے ر کے ہیں۔ 


9 ا ید کے ہے رد بے / 39 ےر 3 845 یاس سر ب کم کے 9 2 

إن كانت قيمة الرهنِ اکٹر فعليه بقدر المضمون وعلى الراهنِ بقدر الزبادة يك لانه امانة في بده 

م 4 سس ری .- سر سط سے ےا3 2 2 و ہے ڈو دے ہچ 2 0 72 دو ص 

دو ي المالك اذ هو کالمودع فيها فلهذا يحون عَلَی الْمَالكء رهد 
م 2 وو_ رر ب و 3 7 


في الاجر ای دَكرنَاه فان الْمَضَمُوْنَ کل تَجبُ عَلی و وَاِنْ گان في فَيْمَة الرّمْي قصل ن 
وَجُوْبَ ذلك ببب الْحَبْسء وَحَقٌ الْعَیْس في الك ابت له قاس ما الجعل انما رمه لَجْل الضمّان 
فَیتقَدر 25 بقذر الْمَضمون. 
رچه: ا تمت زیادہ پوو مان بر بق رش مون 2ل واجب موک اور زاوف کے لر ران داجب ہوک 7 
زاوی مرن کے قض مس ابات ےاوررو زاوا نے کے لیے ے اور زیو یل مت نک ت مان ککا ت ہے کوک ز دل س دہ 
مو کی طرح ہے اس لی زیادکی کاشھنل ما لک پر مو 

اور با ںگھ کی ارت کے علاوہ ج ےم یا نکر کے ٹس ؛کیونکددہ لو رک ابت من راجب ول ے چن کے ری 
کی تمت میں زد ہو ای ل کہا کا وجو ب کی کے بب سے ہے اورک ن ران کے لیے لور ےرک میں اہ ت 
ر اٹل تو ضا نکی وج سے مرنجن بلا زم ہوتا ےلپ اوہ قد رون بی مقر ہوگا۔ 
اللغاث: 

فان مضمون چ شات د ہوا۔ الو د ع ابات دار 
اگمررئن اور ور کی تمت میں تفا وت ہو جت لک اکیا ہگا ؟ 

صورت متلہ ہے س ےک ہلگ رہ نکی ق مت د ن ے زیادہ وشلا و ل TT‏ ست ات و 
( ۰ ) رو پے ولاڈ اک ورت یل مرن بے صرف پاچ و(۵۰۰) رو سیکا تل واجب ہوگااورمشذا اگل ستر (ے) رو پےکا 


ر 


1 023 جلر(۴) SF OX‏ اک یی ® و جن اورک وی کے ا ھکاس مال چا 

مولو ا میں رر ی ہیاک (۵۰)روۓ داجب ہوں کے اور دوسو )۲۰٢(‏ رو هک چول ےی میں (٠)روۓے‏ وہ 
00 پرواجب ہوں گے کوک جب رن نک تمت دین ےذیادہ ہے و مجن پر یق شون یک ل واجب ہوگا اورشال مور 
یس بتز ر مون جوک اج ٭۵۰۰(۶)روے ہیں اس لی مرن 7 ا سو( ۵۰ ) رو ےک ۳2ل واجب ہوگاء اور بای روسو 
)روپ کےسلے میس مرن این اور مود ے اور اگ چہ دو مقددارجھی ای کے قبض بیس ےکن شر لت نے چوک مو اور 
الک کے تی کو ایک می شا کیا .اس لیے اس مقدارکاُنل ما کک ی راہن داجب ہوگا۔ 

۔ وھذا بخلاف الخ یہاں ے ای سوال مقدرکا جاب دیا گیا ے۔ سوال یی ےک طرں لن پد یکی مقدار 
میں کل واج بک ایا ے ای رح قدا درن ھی یس اس پہ مکان تفاق تک کرای داجب ہونا چا سے ادر رک نکیا جومقدارد بن 
سے راد موا یکا کارا ن پر واجب ہونا چا ہے عالالکہآپ نے فو پر اک اے بے چادے مرن کے سرلا د دیا ہےہآخ رای ا کیو ںکیا 
نے آپ نے1 

صاحپ براب ا یکا جواب دتے مو سے فرماتے ہی ںکہ بھائی دیکھوس بکوایک بی وش ے سے اکنا درس تی ہے او رکراے 
او رل کے بب وجوب ےا نزن ے چنان تع لک سبب دجو ب مان ے او رگرا یکا سب وجو بعر نک یں ےاورٹس 
چوک بق د ہیں اور زیاد یکل می مرن کے لیے خابت ہے ال لیے ا پہ پارے رکون کے پور ےکر ےکا لور اکراہے واجب 
موک اور کا سبب چوک ان ہے اوران لب رد بین کی اس داجب ہےء اس ۶ع بھی بت مان اور بتر د ین بی ال بے 
واجب ہوگا اور جوا سے زا ند ہوگا ا یکاک کل راان پر واجپ ہوگا۔ . 
وَمَدَاوَاةً الجرَاحَةٍ وة روح اا امرض وَلْفدَاءُ 7 الْجنَایّة قعل المَضَمُوُن 
وَالّمَاتَة وَالْخرَاجّ على اراهن خاضةء نه من مون لمك والعشر فما يحرج مقَدّم على حَقٍ المُرتهن 
عاق بي ليلل لن في الاقي, لن وَج في لاء بخلاف الإسِْخقَا. 
تنجد: مکا عطارعء چھوڑ ےکی کا عطارعء ام رات کا علا اور جنایہ تک ٹر کون اورامات م ہوگاء اور خ راع اکر 
ران بی پر داجب ہوگا > یوت وہ لی کا پار ے اور پیړاوا دیامن ےت تدم ہکا کیک و ین ران تلق ہرم ہے اور 
اتی یش رین ل یں ہوگا کوکش رکا وجب را نکی لیت کے متا ہیں ہے برغلا ف اشتقاق گے۔ 
ظِمَدَارَاة الجر احةہازنموں ھا دوا_ إمعالجة القرو ح4 چو ںکا علا معا الفداء )ندري تدان ظالمُون )4 
امۇنۃ :مر دار . ۱ ُ 
رژن کے علا نع معا ے وغیرہ کے اخراجات: 
ال عبارت مم کل جن مکل بیان سے کے ہیں جواان شا ءائ شیب دارنپ بیان ممن ےآ پ کے ساس ےآ یں کے ۔ ۱ 


3 ا بل جلرزم) : اون مس ns BEER‏ کے امام دسا جا 

0 ہلا ستل بی ےک اگرعبد رمو نکوٹ مگ جات یا اسے پچوڑے موم ی کون اور مارگ ان بد جاۓ یادہ ےا م 
کر ٹڈیٹ ےت ل وجرسے فدباداءلرنا پڑےلو ا ن تام چزوں س سے ہرای ککا چوضرراورلفت موک وه ران اور م٤ن‏ بلق رمان اور 
مات واجب موا یں خلا مکی جو تست دبین کے برابہ ہوگی ای تمت کے اب سے علاع دمحا اورف یہک صرف مرن پر واجب ے 
ہوا اور جو تمت رن کے امول ا وا سی ےر ب دہ ران اجب ہوگا- 

ندم ستل یی ےک اگ ررائین نے نز ھی نشین کین ٹل ری ہوق اس کاخراج پرےکا لورارا ن پر داجب ہوگا اور من 
اس یس ایک رق بھی نہیں ےچ DAL‏ یکا بارا یی ہے اوردوخراکی ز بین عرف اورصرف راک نک یکھلوک ہے اس 
نے ا کا سی برعا تداورواجب ہوا 

0 تق را تہ یے س ےک ہاگ ار ری وت پی اوا رکا م٤ن‏ ےآ سے مقدم ہوگا چنا یش ربا لے کے بعد ج بے 
ےکا ا ع رین کے پا کیا ےک اورک کے من ےک سے مقدم ہون ےکا وج ےک یش رکانت یں رن سے ہے 
ومن تلق ای ایت سے ہوتا سے اورعی نکانعلق مالیت وا ےکن سے بڑھا ہوتا ےہ اس لے یں وا ےک یکو مالیت 
وا ےن تت د یگئی ے۔ ۰ 

ولاببطل الخ فرماتے ہی ںک راک چمشری ور پیراوار س شیور گیا ہے ت م اس شیو کی ۷۳ے و 
موک کوت بای کش ری ی تن سے اورشر یک کی وچ ےرا ٦‏ نکی کیت سکوی غلل یں ہواء اس لیے ا ںیو کی وج ےلو ر٦‏ 
اف لیس ہوگا کین 1ک کوئی فیس اش مرہو ن میں اخنقا یکا و یکر کے ایا ہن ایی کرد ےلو ای ےکی شیو پیا موگا اور ہے 
خو بطل رن ہوگا کوک ہے ند ےک تت 2 تما کاب نے 
بخلاف الاستحقاق ےا ی۷ یا نگیا ے- 


ت 


ر و کر وور 


رمَا أذَاهُاَحَدُمُمَا ما وَجَبَ علی صاجي تهر کار تاق لَعدممَا اجب علی لأر بائر اقاي 


ہے فا نے وو ق ے 7 کک اپ 
رَجع عليه کان صَاحبة امَر ب بء لان و تل ہیں ہ._۔ پہسنش 
َ‫ لپ ۔ ہے ےدک ا ے ٤د‏ 2 0 او | 

صَاحُة حاضِرا وَانْ گان بأمْر الْقَاضِيٰء وگال ابويوسفت ماي يرجم في الوَجُهي وهي قرع مسال 
9 اوت ' 

الحَجر . والله اعم 


تنجد: اور وو صرق جرا کک اورم ٹن یل ےکی بر واجب تیاور نے ادا کر دیات اوا وکر نے وال لو ر ہے اوردوسرے پے 
داجب ہونے والا وولفقہ جوان شس ےکی نے تی ےم سے خر کیا وہ دوسرے سے وائیل لٹ ےگاء او می ایا ہگ گوی کا 
ےی نے بی اے انفا کا کم دیا تھا اس س ےک تاش کی ولایت عام سے جخرت امام ابوحفیفہ ولچ سے مرو ہ ےک ہاگ رخر چھ 
کر سے وا ل ےکا ای موجودہوتذ وو ای سے واب نیس لے سکم ہر چند برانفاق ای کم سے ہو امام ابو لیسٹف واو فرماتے ہیں 
کک دوٹوں صورنوں شس واہں کر ہے اور یسل تچ 207 ے۔والترا 2 


لیے جلر(م) O‏ >0 کر DE‏ کو رن اورک وی کے اکا وای 
ران کی ای ککی طرف سے خی رو اجب اخراحجاتگ اح : 

ال سے پیل ہے با تآ یی س ےک طفاظت اور اصلاع کے جوا سے سے و جوب فق بی ران اور مر نکا عم الیک الیک ے 
چنا نات کے مما رف مرن کے ذمہ ہیں اور اصلاح ہے تاق جملہمصارف را جن پر واجب ہیں اب اگ راہ کی جنات کا مکا 
سرن ادا کر دے ما نکی اصلا یکا م یش چو خر کرد ےلو سب سے ا یرد یھا جات گا کہ دائن اور م٤ن‏ نے ماوجب 
عليه کے لاوم جوخر کیا E SE‏ سے با لوں تی اپی خوش وی سکیا سے اکر دو ری 
صورت موسق اس الفاق می دوسرے رای اورقاش یکا جک شائل نہ ہوتب لو ےبرح او روح مھا جا ئۓ گا اور لارجوع فی 
البرعات ق ون ر وا کو ی ےا ووا کا ہیں موا 

اور ار بی صورت ہو شی دوسر ےکا بب اتقات خود ای کے ا قاشی ےکم سے ہو اس سورت میس اسے این ای تخ 
واہں لک ن ہوگاء اس لی کار ای نے ہی اننا یکا دیا اقام ےک و وا یکووا لہ کر ےکا ودار ہوگا اور اگ رت شی 
ےکم سے اس نے ری کیا ہوگا بھی اسے وائیں ےکا کن ہوگا کون تی کی ولا یت عام سے اود ال اعم د ینا دوسرے ای 
ےمد سی ےکی طرحع سے ء نر اس صورت مم ںبھی وای ضروری ہوگی۔ 

وعن ابی حنیفة معز الخ ا کا اسل ہہ ےک ارال ایی یں توکسی طرع کاکوئی اشتلافنییں سے لیکن نوادر بش 
امام صا حب شوہ اورامام ابو لوست تھی کا اف کور سے مس کی نوحیت ہے ےکم دا من اورھنمن میں سے تھے 
طرف ے ٹر کیا ہرگ ا کیم جودگی یں شر کیا ہوگا او وہ اس ے واب یں نے سا واو اس نے ی ےم 
سے تی کیوں رغ کیا ہوہ ہے تیل امام ااوعطیفہ وی کے یہاں سے ابام ابو لیسف ای کے یہاں خر کر نے دالا ب ورت 
دوسرے سای سے وائیں سے کا سے خواہ دوسر ےکی مو ودکی یس اس نے خر کیا ہوا کی مرم مو جو دکی میں اور ست سیل م 
یں ب0 بے ازا :اق اور با لغ تاوا کی موجودگی یں کور قر ارد ے دےاو ےکر قز اور 
برک ہوگا اور تحقرات صا ان چنا کے بیہاں تم ہوگاء اکی طرح ورت مستلہ میں کی دوصرے سا یکی موجودگی میں اکر کی 
نے خر کیا ہت اکر چ ہہ اناق تاش کی اجازت سے موک امام نشم لٹ کے یہاں دوسر ےکی مو جو وی کی وج ے اتی ےکم 
ادد ای کی اجاز تک اتپا یں ہوگا اس لف کوخ یج کی ہوک رتم وایکں لی کا عم ہوگاء اور عراست صاع کے یہی دوسرے 
نی اس مو جور ی ک کو اتپا رکیں ے, اس لے اض یکا کم موشر ہوک اور ا کی ولایت کے عام ہو کے کی وجرے دوسر ےی 
خر کرنے وا نے اش کوواپیں لی کات نیس ہوگا۔ 


44-4 


باپ مَايَتو تاه اتان به ومَالايچۇ 


٠ ٠4 


یہ باب ان چززوں کے بیان یش ہے جن کا رشن لا اور 
ین کے گوس ران ینا ہا ہے اور انز یں سے 


ال سے پیل رہن اورمق مات رآ نکااجھائی بیان تھا اوراب یہاں سے ا نکی بیان ےا اور اہر ےک امال کے بعد 
لصيل ا ا ےت ما تن اما کس 


و روو ووو ر ب لے ر9 َ ۶ 
گال ولایجوز رهن الماع ء قال الشَافمی ماد جوز وَلنا فيه وجهان أَحَدمُعَا بتي على حُکم 
ہے سے ق دے کو کرو ہی یت ث_ و دوم 


و مرو لب سج و یی رعنده المّشَاغ يقل 


دھطھ لی ے 


هو الْحْکُمْ نه وهو تنه ليم > الثاني ا وجب بے سم بت لاه لم یشرع الا 
ڑم با از باقر إلى صر م وهر الا من الرجه الّذیٰ ناه هكل فلك لن بالدَرَام 


E PE 


ولايفصي إل إلا إِسْيِحْقَاق الْحَبْسء جوزتا في السُمَاع يفوت الذَرَام لته لاب مِنَ الْمَهابَاة فيَصِیْرٌ 


تر دج بے ے ETE E‏ 


گا ا5ا قال رَهَنتك يرما وَيوْمًّا لاء رھدا يجوز فيما تمل الْقَسَمَة وَمَالایحتیلھا. 
تنجہ: فرماتے ہہ کشت رک رکو رن دنا ہا ہےء امام شاق ول ہے ہی کہ ہار ہے اورا سے ٹیس جماری دو 
یں ہیں: 

() ان می سے کی رجن کم پپنی ہے یوگ ہوارے یہاں رہ نککا گم ہی استیماءکا جوت سے اور یےاکی رش 
شور یں ے -ے قد شال ہواوردومشاغ ہو اور اہم شاق ولچ کے یہاں ما اس چ وتو لکرت ہے جوان کے بیہاں را کا 
م ہے اور ودا کا ئن کے لیے صن بہونا ے۔ 

(۳) دو سرک وکل ىہ ےکم رش نکا موج یں وام کیو رہن تیش م وکر ہی شرو ہوا سے پا تو کی وج سے یا 
توو رہ کی طر فنظظرکرتے ہوۓ اور وہ اط ر لے کے مطابق مضبوٹی ماک ل کنا سے ےکم جیا نکر کے ہیں اور یسب امور _ 
دوام ےل میں او رحس روا مکی طرف ظا جس یی ہو ے اور اکر م مشا یش رہ نکو چائز قر ارد ے دی ںو ووام 
اوت ہو جا ۓگا یوک نع ٹیم ضروری ہے نذ ہے ایا ہو جات گا کگو اک دا جن نے ہو ہا س ے ایک دنکھہادرے پا 


7 الہاے جلر(۴) E DHOR‏ ران او کرد ام واگ ٤‏ 
رن درکھا اور ایک دن یں رکھا ایی سان چ وں یش رن پاس سے ہنی کا اتال کی ہیں اوران می بھی چائ نہیں کن جو 
کا ای یں رکتیں۔ 
اللَاتُ: 
«[المشاع پچ سر ترکہ۔ ہایبتنی 4 یاد ضا ے۔ طالاستیفاء ) صو لکرن-۔ داتقعیین 4 کن ہنا و الڈوام مہ پیش 
رہنا۔ المھایاۃ دفو ںی قم ہاری باری۔ 
مشار کا ران اددام شاق و کا ا خلا ف: 

و رٹ کل یہ ےک ہمارے کل ۲ ہے لجاز رن کے مہو نک ا 
وی شد ہو ضروری اودلا زی ہے اس کے خلاف اماق و کے یہاں فارع ران چان ےخواء 2ے جم شدہہو پات ہو 
دراک ل اس اختا فک وج رن مم اختلاف ہے جار ےن بک مشا اور ینیم شدہ زی اس کا کر ین ہے٤‏ اور 
اس لے مشائ کا رہ بھی جا یں ہے اس کے برغلا ف امام شال ول ھی کے یہاں کک مکی مرہو کا کے لیے تین ہونا 
شی تی کے قائل ہونا ہے اود مار اورشترک چ رکوک فر وخر کیا جاسکنا ہے اس لیے ا کا رہل نی ان کے بیہاں ہار ہے۔ 

والغانی الخ مشا کے رن کے عدم جوا پہ یہ مارک وکل سے کا حاصسل ىہ ےکر نکا مو جب دای کول ہہونا ےہ 
کوک رین متروش ہوک ی شرو ہےء ی و سق ری فرہان مقبوضة کی وجرسے یا پچ رن کےمفقصسودکی وج ے لڑقی رن سے 
اتما میتی اورا موی حاصل ہو جا ےک راہن رک کار کر کے پرا رای کے مو جب اورمتقصد کے مطا لی ال کا دای طور 
مجن کے پا لبیل موتا شرط سے او یجس وای ای وقت مال ہوگا جب رن ایآ د کی کیت ٹیل ہو اورا سکس یکا 
اراک نو ای ےم کے ہی سک مشار کا رجن جا نہیں ہے کیو اکر ہم مشا کے رن نکو چا دراد ےد یں کے مہایات 
یی موان کشم لا مال مرگ اشن مر مون ایک دن کون کے پا کی رد ےکی تو دورے دن دوسر ےش رک کے الد ےگی اور 
رن نکا مو ج ب کی پل ہو ہا ےک اور ایکا مق کی فوت ہو جا ثئ گا اور مایا ”جا ےگا کے داہن نے من سے او ںکہا ہوک 
رهنتك یوما ویوما لا ٹل نے ایک دن تر ے پاس رہن درکھا اود ایک دا نیل رکھاء تلا ہر ےک اس ورت بیس رہن گی 
ہے اس لیے سورت ستل می بھی پوت رہن مشا میس مکی بات لی ہے اس لے اس سورت بھی رن اگل اور غر چا ےء 
اور یی شد ہچ ڑکا رجن چا ہیں ےخواہ اس ںیما احا ل ہو بات ہو۔ 
بخلاف اله حي تجوز فيم فيا ايحتل القَسْمَة لن المَاع في هة عرامة اسم وهو فما يقم ما حم 


ور ۶ د 


لهب املك وَاْمُمًا ع يقل وههنا الحكم فوت يد الإستيقاء وَالْمَُا ع ليب ران گان يحمل الْقْسْمَة, 


تر چہ: رخلاف ہے چان ہہ زی وی مھ ۱ضا ل نہیں ٹیس ان میں مشاع کہ جائز سے ؛کیوک نی مک وان ہہ سے 
مامح ہوتا ہے اور ےا چیزوں مم ہوتا سے مج نک ایم ہوکتی سےء ر ہا ہیک کم تو دوییت سے اور مشار علکی تکوقیو لکرم ہے اور 


0 بل ہلر) TA ED 0 ٤‏ ® و رین او رکروئی کےا انل چا 


یہاں (ررن س )م راتفا وکا وت ہے اورمشا ئا ےق لی سکرتا اگ چو نی کا اتال ترس ہو ۱ 


مثا کے ہہب کا ماوروچہ: 


ورت کلم ہے س کہ ہی ہکا رن ے للف اور الک سے چنا اکرو چ شک ہوکیں وتم ےق ی ت موو ا کا رک 
اچ ہا یں این ا کاہبدرست اد جائ کو مشا کے ہیر ھار ےک نادان چ ادر فار ےکی کا وان 
و ں اح ےک جا ں تمم اال ہو کن جہاں مک اتال ن ہووہاں ہے مان مکش ہدگا E E‏ ہی سکرو مشا جس 
س تیمک رخال نہ ہوا یک ہی جائتز ہے اک لی ےکہ ہکا م کیم کا موت ہے اور مشار موتا ای سے مان یں سے بلمہ مشاع 
بھی کی تکوتبو لکرتا ےہ اس لے وہ مشاع جوش مک ال نہ رکا ہو اک یا ی کے مان ران ب کے پک 
پراسمیفا کا خھدت ہے اور مشار ال سے ماع ہے اس لیے مشا یک رع رت ناج ےخواہ ای می تیمک اتال ہو یا ہو۔ 


رلا یَجور مِن شریکہ؛ نه لابقبل حُکمَة حم عَلی الوَجُہ الوَلء وَعَلی وجه الثاني سكن وما کم املك 
یوما بحکم الرهن فيصر کان رهن يَوما وَیَوما لا 
رچه: اور اپنے ریک کے پاک ےکی مشفا کا رہن چا ہیں ہے »کیو بی وسل کے مطابیق مشا ا ے تو لیو کر ےکا 
اوردوسری ول کے مطابقی ایک دن ووم ایوس ر ےک اور دووسرے رن کم ارا کول ےگا لڑےایا ہو جات گوگ 
ای نے ایک دن ران رکھااورایک دنک رکھا۔ 
رک پاک رک دکھوانا: 

صورت متلہ ہے س کہ مشا ‏ کا رن د ربک کے پام درست سے اور ن بی اش یک کے پاتجھ درست 2-200 
رک ماع کے مرم جوا زک دوڈیٹیں میا ن یک ہیں : 

0 ال سے یر استیفا ءکاشجوت یس ہوگا جو راکم ۔ 

O‏ ورس دائ یکا جوت یں ہوگا جورم کا مو جب ے۔ 

اور ہے دوٹوں ہیں جنس طرع غی رش رک کے پا مشا )کو رہن کے میس فاہت ہوکی ہیں ای طرں خودشریک کے پا 
1ء َ0 * چنانی کی مل نو اط ری خابت موک یکم مشار کے ران سے ید استیفا کا شوت تی 
نیس ہوگا عالاتگ ےکک گم ا کے مطالقی رن چائ ہیں ہوگا اور ای طرح ول انی و 
ہا ہیں موک ءکیونکہ رہ کا مو جب ومقص یس 7 ے اور اں سس دای فوت سے بای یک جب عرقن یش ری ےلو 
ایک دنم ہون ال کش ری ہو نے اورنص ف کہا تک ہو نے کے تیار سے اس کے پا یکو ہوک اور دوسرے دن شی مرہون 
تیار رہ کد ر ےک اود میک دن من رسک او رای دن نہ رسک ےکی طرح ہے اور بیصورت نا جات سے او رای زا ریک کت انس 
مشا کو رک درکھنا ھی نا ہار ے۔ 


انال بر0 LN DEIR‏ ھکر کت 


والشَيوع الطَّارِي بَ مم اء الرهْنِ في رِوَاية الَصُلِء وَعَن أبي رسف رماي انه انم لان حكم اء 
اسل من ن حکم الاعداء فَاشْبَة ٤‏ الهبَة. 
ج ˆ` 
ترچه : اورشییو رع طاری سوط کے مطاب با ئۓ ر٠‏ لور وکنا ہے اور امام الو لوف ول سے قول ےکک ر ہکم یوک بتاک 
م ابتقراء ےم س ےآ سان ے٢‏ اپاپ کے مشاب ہوگیا۔ 
اللغاث: 

الطار ی ب عا سی ہو ری ۔ ر سل یاد ہآ مان ۔ 
عارضشی شیو کم : 

چو طا رک سے مراد ہے ےک مر ہون می بترا کی ککاا تا قی یں تی کان بعد میں اس می ا خقاق طا ری اور پیا موی 
ہو شوج طا ری کا م ہے س ےک وط مل اسے ما بقاسے رن قر ارو کی ےی اکر چ ران چائز م وکر عقر ہوا موک شوخ 
طار یل وجہ سے اس برفسادطارکی ہو جا ۓگا- 

وط کے برخلاف امام اب ولوف بھی سے منقول ‏ کے ابتدائی وم تو مفسید رن ہے نان یشیوم طا ری مشیر دربن 
یں ہے مکیوکلہ بقا ءکا عم ابنقراء ےم ےآ ران ہوتا ہے اور بقاء مہو او رنخفیف ز پادہ ہو لی ہےەاو رج یط رح شیو طا ری 
سے ہبہ فاسداور با لیس وتا ای ط رع من مکی انل س ےکوی اٹ کی بڑےگا۔ 


rp $8 


NOG E 5‏ ا وی صا وی کے پور رہ مور ٌ 
وجه الأول ان الإمتناع لِعَدم المحلية وَمَايرجع ! اليه فالإبعداء والبقاء سواء كَالْمَحرَمِیة في باب النگاح» 


بل لهت لن الْمْشَاع يقل حَکمَه مین > راعتار اض في الإبدَاءِ تفي العامة على مَا 


3 سے ور دو ےد 


ينا وَلاحَاجَة إلى عار في حَالة اء رَلهذا يصح الرجُوع في عض الهَة ولايَجوز فسخ الد في 
تن جہ: تول او لکی دل ہے س ےک رین مقار ک متو ہوناتحلیبیں کے معدوم ہو نے اور جھ یگ لکی طرف رات ےا کے نہ 
ہو ےکی دج سے ہے لہا اقراء اود بقاء دولوں برابر ہو کی کے باب کا می شف رعیت سے برخلاف ہہ کے ءکیوکا مشا اک م 
Ty 7‏ ہت 
پل اور عالت بقا ویش فجن ہکا انارک ن ےک یکوئی ضرورتننیں ہے ای لے ٹن ہبہ مم رجو چ ےلیک نٹنتضش رین می فت 

پا یں ے۔ 

اللغاث: 


8 الامتنا ع ٠‏ انا« المحلية ل مون ل ہوا ا المحرهية کرم ہونا۔ 


7 001 ہلر(م) AIL DENGE ULATED‏ ۲ 
ماورہ سک وضا حت اور وج: 
امام ویو نے مس وط میس شیو اوعفر رہن قر ار دیا ہے ا عیارت میس ا یکی ول با نک یکی سے مم کا سل 
بی ےک مشا یش ئن بن ےکی صلاحیت تی کی ے کوک ای می لیت معدوم ے او رں چرس لیت ہی تہہواس میں ابتراء 
00 سے کے باب کا ل ریت جح ےک لگارت سے مکاح ام سے اس میں اترام اور بقاء 
دووں حوالوں سے اور دولوں حالتول میں ترام ے چنا شیا نی فیس زی کی وو ازفا 2و9 ھ2 
ا س کا عم موتو تفر بی اجب سے یوت نس ط رح ابتداء رضاگی بن سے کا حکرنا ام سے اک طرع بقع کی کرام ہے کوک 
رضا ی کن کیت تکارت کی معدوم ہے ای طرں متا می ںی رن مدوم ے لا اہتزاء اور بقاء دولوں می ےت 
عالت می مشا کا رن انیل ہوگا۔ 
بخلاف الهبة الخ فر مات ہی کہ کا مگ رین سے الک اور جدا ے اورشیوع طا ری ہبہ کے لیے نعل اورمش یں 
س لبون مشا ہبہ ک ےگ می ایر تک وق لکرتا ے او رکم کا تیو کر نا ی اس کے جوا زکی وکل ہےء لپا ا سے نےک راتا کنا 
زیت مان ہے۔ 
واعتبار القبض الخ اک ا کی ہہ ےک ج بآ پ کے بیہاں شیو ج طا ری سے ہبہ پان لیس موتا و آ پکو چا س کے 
تام قسمت چیزوں میس ابتداء کی ہبہ جائ ہونا چا سے اور تعض یرہ کی تی رک ای جا ہے صاحب کتاب ای کا جواب د ہے 
ہو فرماتے ہی کی کم نے ابتداء جو تم ہکااختبا رکیا سے وہ اس ل کیا ےک وا ہب رکس تکا وان ٤‏ ئپ 
سے پل جا ؛کیوکدداہب نے صرف ہکا اراد ہکیا ےم کے جاوا نکا اراو اور ات ام نمی کیا ے اک لیے کم نے ابتقداع زیو 
مشرو طقر اردیا ے اور چوک قاع قسمت اشیاء س تتن موک اس لے ابتراء مقا ق ل تسس کا ہبہ جا یں ہوگا اس کے 
برقلاف عالت بقاء ٹس چوک ےکوی رورس ری او راس صورت می واہب تح تک تاوا بھی واج ب کیں ہوک بنا 
عالت بقاء یل مشا کا ہب ان سے گر ہویم کے قابل ب یکیوں ہو ای E‏ ےک ہے 
دجو حکرنا ی ے لی نے کوک یکیت کیا ای کے بعسنہ پیا أ گا نے کے لیے ا کیت میں سےکھوڑ ا سما حص 
واب ےا تو ای سے کٹ ہبہ ےکوی اث ریش ہوگا کیہ شیو ری طا ری ے جوشیطل 2 ا برقلا فا ار یش 
رک میس پا جات اور راہ کیت کا ہج حصہ وائیل نے نے تو رک ہاگ ہو چاے کا ءکیونکہ رہن بس طرں شیو ہنا سے 
بی وجا تا ےا کی رح شیو ری طا ری ےکی پل ہو جات سے۔ 


قال وَلَارَهُنْ تَمَرٍَ على روس ال نخر دون لتحيل ولا زع الذرْض دُوْنَ رض ارهن اليل في 
وت ¢ E2‏ ار سے 
رض دوتهاء لن ورپ سس ےت رگا اذا رَهَنَ 


رض دو النخيل أو ُو الع أو الیل دون لمر ن النْضان يرم بالطَرقَیْ فَصَار اَصل أو 


أ جرم ہر ہیں is n BERIN‏ 


امرون ذا گان ابماس بِمَرْھُونِ لم بجر ته يمك قب الرَهْيٍ وَخْذۂ وَعَن أبي حييفة 
علیہ أن رهن اض بون الجر جايو ن الجر سم ابت فيكو ياء اجار رهه 
بعلافِ مادا رَهَنَ الڈَارَ دون البَاءء ون اک اسم للمبلى فيَصِير راه جَمیع رض رهي مشغولة 
بولك اراهن ولو هَن ول بِمَوَاضِعهَا جار ن هزم مُجَاوَرة وهي اتمم الصَحة. 
تنجد: فرمات ہی ںک ورخڑں مو ج ولو ںکودرض3ں کے بخ ر ران رکھنا ہا ہکا سے رتو AE‏ 
رکھنا ہا ے اور نہ ہی زین کے بی راس میں موجوددرضنز کا رہن چات ےء اس لی ےکم رہون اس یز ےل ہو ے جو لتق 
رمو ن کی ہونی لپا رشا ت کے ی یس وکیا ادرا ےی ,2,۰ کو رن ا ےی کان 
رھ ا یک کو چو کر ورخ کو رہن رکا ءکیونکہ اتصال طرش سے تام ہوتا ہے تو ضابطہ ےہ اکہاگرمرہون ایک یز سے صعمل ہوجو 
مر مون نہ مولو یہ چان ینیل ےکن تھا عون بر کر نامک نہیں نان 

حخرت امام ابوحیفہ ٹیڈ ے مر وک ےک درخت ےکر نکارئکن جات سے کوت ددشت ا گے وای یکا نام ےہا 
درخ ت کا ا لکی چک ہحبیت اشام ہو جا ےگا اس کے برخلاف اگ ری نے کارت کے عطادہ دارکو رہن رکھا (تة چا نیل ے )کیو 
نای کا نام ےن ہے اورک زج وکن رک والا وکا حال اک وہ رام نکی ایت کے سراتھومشخول ہے ء او گر ورخ ںکوا نکی مہ 
یت ران رکھا ق چا ے یوگ ادرت ے اورعمادرتعححمت رن سے ما یں ہے۔ 
اللغاث: 

الشائع ک بھیلا ہوا مشت کہ بإ النخیل 4 و رک درشت۔ بجاو رة پا ی پاک ہونے وانے_ 

چ ےک ج وک طور سے رن رکھنا: 

ا لک عبارت مم لن سل یان کیے گے ہیں۔ 

0 اکر مر مون رم مون سے اس طرج شط او مل ہوک ا اط کے لی تما م مون برک رن کن نہ مونو ای صورت 
یس رہن جا ہکس موک یوت ہہ مشار کے ور سے میس ہوگا اور مشا ع کے علق ری وضاحت کے ساتھ ہے با تآ چیہ ےکا کا 
7-- ,0+4 

خلا درشت ے اور ای ريل گے ہوۓ ہیں نو چلوں کے بر درخ ت کا ران جا نہیں ہے اک ط رح درخت خر 
چاو کا رکن چائزنیس ےہ زین می یھی گی ہے لاکن کے بیز می کا رن چا کا ہےء ای ط رح اک رز ین میں درشت 
گے ہیں و درضنوں کے خی زا کا رک جا ہکا سے کموک ان ٹس سے ریک سورت بی مرہون خی رمرہون کے ساھ پید ای 
طور رتل ے اور اتا ط کے اقی تھا مرہون ب ن کر نکیل ہے اس لیے مہ مشاع کے رہ نکی ط ررح مدکی اور مشار کا رک 
جات زی لزا ان عصورقوں یں سے کی کی صورت نیل ران ایی ہے۔ 


9 ہے ر DP IER‏ ین کر رن اورکر وی کے اجک وم ای ( 

و کذا إذا الخ ا کا اگل ہے س ےک طط رح کل درشت سےصعمل موتا ےق ز کن ےل رہتی سے اور ورای 
زین سے جڑے اور گے ہوتے ہیں ای ط رع درخ کی بک ےل ہوتا سے اورز میں کی یس مشغول رہق ے اپ زا یط رفین 
سے اتعمال ہوگا اوراوردوفو ں طرف ے بب اتصال جواز رن ے ال ہوگا_ 

0 وعن أبي حنيفة تل ا کا ای یی ےکہقاعد ولیہ رورو سے اسیا کر تے ہو ےن بن زین نے امام انم 
5 ای 0 و ا ت یا ےک 
کا نام ہے اہ ذایے الا وچا ےک کہ دان نے درخ ںکوا نکی جکہوں میت رہن سے ال کفکردیا سے اور اس سورت ٹیس چوک تھا 
تب ہے اوردرخضتز کی وج ےکوی ع ڑ اورا نیش ہوگا ءال لے ریصورت چات موی _ 

اس کے برقلا ف اگ ری ےک راورن رکھا اورا کی مار کو کک سے ی کرویا یہ جا نزیس سے یوک دنا اورقارت 
اس چک نام ہے ت کن بے ہنی گیا ہے او راس بنا وکوز جن سے ا کبھ یی سکیا چاسکتاء ال لیے پیا ہ ےگو را جن نے 
انی ری زن دک کدی ہکان چوک وہ ز بین اب یبھی ا سک کیت کک بنا کے تھ شخول ہے اس لیے بیہمشا مع کا جن ہوا 
اورآ پکومعلوم ےکمشا )کا رہن جا یں ے۔ 

0 ولو رهن الخ رت کن ا ضس کک ن رن ن و 
اور چا ہے یوت زینو ں میت رہن رکھنا مجادرت اور وی ے اور جاور تک رک ہے ا ہے کوت ای میس جرح 
تی شیو میس پیا جاتا۔ 

ہے ہو 


a‏ و oc‏ 7 گر گے 9 ٦‏ کر و سے 2 کے کی کد رد 
ولو كانَ فيه تمر يَدخل في الرهنِرلانة تاب ع لاتصاله به فيدذخل تبعا تصجيحًاللعَقدء بخلافِ البیعء لان بیع 


الل ِدُون المرٍ جائ ولضْرورة إلى اله من عير رہ وَبتعلافِ الَا ع في الذارِ عَيْث لَابَدْخَلُ 
في هن الا من عير کر نليس بابي ِوَجُو ٿا وَگذا يذل الررَ ع وَالرَبة في رهن الارْضِ وَلابدْحُلُ 
کت دو ا 
ر : اوراگرورشتم ی9۶۶ ۳۷ئ0 ےکا مہ کوت درشت ان ےل ہے با 
عق رکچ کرنے TNs‏ قل 7 برغلاف ع کے وک وت کے خی ھی درو ںکی جامڑے اورصراحت 
کا ورو ںا بین دا لکن ےک یکی روز ٹین اور غلا فک کے ما مان کے ا و سرحت کے ات ضائا نب کر 
کے رن میں دا لیس ہوک کیرک ماما نک کی طرع جا نیس ہے ءادرا لیے ہی زین کے رن می یتیاور یم دا ہو انم کی 
ین ئ داھکی نیس ہو ںکی اس و لکی وج ہے کے مکچھوں کے تلق یا نکر بے یں ۔ 
نمر و کی ہوئی۔ مالدخیل ورک وشل وال طبة 4 تابد العم رة ال ۔ 


9 آ الہاے جلیر9(م) و SEERA‏ رن اورگروٹی کے ا کام ومرائل ۹ ۱ 

ما گی ئن اوران یں فرقی: ٰ 

ای عبار تکا مق بج اور ران کے دورما ن فرق کی وضاح تکرنا ۶ ا ےکوٹی ورک 
رک رکھا اور ای میں کچل گے ہو سے ہیں فے چوتلہ درخت ان چلوں سے اور کچل درشت ےل میں اس ے اس کے ماخ 
ہوں گے اورعقد رک نکچ کر نے کے لیے رن میں ول جہوں گے مکی وک اگ رو ںکور٘ن سے سی قر ار دی ہا ےکا تو شا کا 
ران ہہوگا اورا پ پڑھج ہی ںکہمشا کا 7-0 ےت 

ان ات ا و وت 7 ہے اورا میس موچ دلو ںکوکیس جیا تو بل جائع ی نکر بی میں قل 
نیس ہوں کے ءکیوکمہ ہا ںچھلوں کے بخ بھی عت ر ہو اح ہے بجاو بصراحت ےن یلو ںاوخ کن ا 

وبخلاف المتاع الخ ا کا عا ل ىہ ےک ای نے انا گھ رر رکھا اور ای میں پوس مان تھا رمن مر کر 
بوک کا سا مان رن یس داش اور لی ہوگا کیرک لاع ہونے کی ور ےک عقر کے یش نظردرشت کے رہن میس شای 
کیا کیا ہے اورسا مان بھی ط رع س ےگھ کے تا نیس موتا ال لیے سامان صراحت کے رن می دقل شال یل ہوگا۔ 

وکذا یدخل الخ فرہاتۓ ہی سکرس یٹس نے زین رن ری اور ای می کیک یھی بای کی او رو ںکوھلانے دال 
ھا کی ی یدددفوں زی چکگ ز ین کے ابع اور ای سے مل ہیں اس لیے زین کے اتی اح رای مس دال ہو جا نی ںگی ‏ 
من ن یس برو صراحت اور وضاحت دالا مو ںکی کیرک ہب جس ان 082-071 ہے اوران کے لخ بھی بیع عقر اور 
درست ہو جات ۓےگیا۔ 


کے رج 


َيل البناءُ والغرس فی رهن الارّض والڈار وَالْقريةلمَا دگرناء وَلَو رَه الذَار بَا فيه کا 
ترنجد: : زین راو رگا ول کے رن ٹل کارت اور لود ے واشل جہوں گے ای رم لکی وج سے سے ہم یا نکر کے ہیں اور گر 
سامان می تک کو رہن رکھا تق چان سے ۔ 
اللََاتٌ: 
الہناء بیکارت بلک ۔ بإالغر س پچ لودے درشت۔ 

کی رین: 

ورت متلہ ہے ےک اگ یخس نے زان کن کی با یکین رکھا اگ کول رن رکھا تو ای ران شس مارت اور اپد سے 
یرہ جو اس ز جن مکان او رگا ڑں یش ہوں گے سب داقل ہہوں گے کیوکہ ہے چم کی ز مین ویره کے اع اوران سے تمل 
ول ل ہیں اور عقد کے لیے رن مس شل ہو ہیں٠‏ اور اگ کی ےگ رہن درکھا اورک کے سات مھ ا کا مسا ما کی رح 
رکعد ی اورساما نکی وضاح کروی بھی رجن چا ہوگا یوک کو یبھی چ ماع ہک ے۔ 


وو ون 


ا 7ے 7 7 9 وو 6 ت 
7 استحق بَعْصَة اِنْ گان ِي يجوز ِء ارهن ليه وَحْدَۂ بهي رھنا بحصته وَالا بطل كَلَهء لان 


7 023 جلر(م) BEER XETER‏ رین او کرد LOE‏ 


وو 


الرّھْنَ جُعلَ كانه ما وَرَد الا عَلّى البَاقي. 
تنجد: رت و ھت سو ےش 
اق رےگاء ودنہ ورا رن پاش مو چا ۓگ ہوک رم ایا خا کیا ا ےک اگوی اک ود بای ے بی ہواے- 
ارش رہ ںی اورا کل ےا م: 

سے ےی و ا ا کس نے نف ا 
اکر بای مکان ب ز می نکی الست ای م رک ابنتقراء ا کو رہن دکھا اکتا موت اس اتاق سے رہن اع لیس ہوک اور ای مق رار س 
رک بال ےگ اور اتاق کے بعد لو ںکہا جا ےگ اک ابتراء ھی سے بای برک مضحقد ہوا تھا اور گر اتاق کے بعد ای ز کن یا 
مکان کی مالیت اتی ہ وک اسے ابت اء رہن تہ رکا چا کا ہو اس صورت میس پرا رہن پل ہو جات گا۔ 


وَيمتع الس کون الٗاھن أو ماع فی الذار المَرَهَوْنَة ركذا مَتَاعَ فی ال رعَاءٍ ال رت نے 
صن و ِي ر المرهونو ر في رون ویمنع ت 
ٹ ووو رار ےر وا وو 


الدَائة الْمَرْهُوْنَة الْحمْل غَلیْقَ قاد ي تی يقي الْجِمْلء نه شَاغل لاء ا ا رق سز 


ا 
2 ۔ اسر مر مر سے سی می سے وا 


حیث د و رَه تاا ا قا إل لن الله مَسْهوَة به فصر ما إا رهن ماعا في دار و 


سے سے سے سر ا 


لار رالغاي بعلافِ مَااذا زورک ل کا یم ی یه زع 68ج کر عب 


ب Ld‏ م۴ ۵ E‏ ا ك3 ص 
یت ایکون هنا تی نزع نها کم يسمه اليه له ن ترابع الدائة رة المرَة لخي حتى 
دحل فمن عَیْر 


3 


رچه: اور وار مر مو می رام نک ا ای کے ساما نک ہونا یم ے اٹ ےاورا لیے ہی مرمون بن ںی ساما نکا مون( کی 
ا تم ے ) اورداب مرمونہ پر بو کا مون کی تیم سے با ہےءاہداج بتک دابہ یو اوا ر تہ د ے اس وق تک ک لیم تام یں 
ہوگی کیرک إو ج چو پا ۓےکومشخو لکرنے والا ےہ برخلاف ا صورت کے جب صرف بو چ کو رہن رکھا ہک چھ ات ےک چنا چ رن 
تام وگ جب چو پا رمن دا ئک کدی سے کیوتگ داہہ بو تھ کے سا توم شخول ر ےگا او ایی وکیا کی ےک شش سا مان رک مایا تن 
یس سا مان رین درکھا اوک اور بن یکو رہل نکیل رکھا۔ 

اور برقلاف ال صصورت کے جب سوارگی رعو جود زر نلو رک رکھا یا اس کے س می موجود لگا مکو رن درکھا اور ز بین اور لام 
کے سا تد سوا رگ یکو دید یا کا ہگ ہا لک کہ را کن ز کو دای سے ال کہ ے اسے کن کے جوا کرد ے »وگ ہے 
سے بے یت E‏ ات ئ سد کت 
متو بیس اقل ہو جا گا۔ 


و OER SBS OS Sr ai‏ ین او کرد کے کا و سال چ 
اللغاث: 

واتسلیم برد واس ےکرا۔ ب[شاغل خو لکرنے والا۔ اعا متں۔ سر4 پلان۔ ام پہ 
ام ینز ع ا کوک ہر نے تو ابع ۲4 de‏ 
را اگ رمشقول ہوؤ ورس یں : 

ورت متلہ یہ ےک عت رہن ای وقت تام اوزل ہوک ج ہی رکون باک فش ہو ہا سے اورمرہون 2-1 
طبر سے راج نکاکوئی اویل بال در ہے می دج ےکی مرہون یس را نکا سامان ہو یا ودرا سم ہو مریہون می صلیم 
یں موک اہی ی اک رم رہون بن با یگ اورتھلا وغیرہ اور ای میں راب نکاس مان موت بھی لیے تق نہیں ہوگی ای طرح 
اگ ری ن ےکھوڑ رن رکھا اورا ی برا کا سا مان لہا ہوا ہو کی لی تق ق یں موی ؛کیوکہ ان تما صورتوں سم شی مرون ران 
کے کے ت ر شفول سے ج بک کی ران کے لیے رمو ن کارا کے کت اورترف سے پاک ہونا ضرورک ہے ای لیے . 
ج بت کگھوڑا او چ پا دا نکا سامان اتارضددے اس وق ت تک لیم ج میس موی _ 

اس کے برخلاف اگ رس ینس نے صرف چو پا یکا سا مان دنن رکھا ادر چو پا یکورئ نیش رکھا تو جب و وکھوڑاسا مان لا کر 
من کے پا س کیچ ہا ےک و تلقن ہوجاۓےگی کیہ اس سورت میں مہو کی کے جن کے تیر شخو لیس ے۔ پک خوو 
مرہون کے ساتھھ دوسربی چیہ شخول ے ج ومک لیم او رف لیم کے لیے ماع ٹنیس ہےاور یہایس بی ہے تی سی ن ےگ ریا ت 
یش مو جودسامان ران رکھا اورک راور بت کور ٹنیس رکھا و بھی لی تق ہو جات ےکی اورم یہو نکامگکھ ریا بن کے ساتوہمشخول ہو 
کت تی کے ان یے۔ ۱ 

بخلاف ما إذا رهن سرجا الخ فرماتے ہی ںک اکر کی تی نےگھوڑے ےکی مو زین یا ای کے سر کی ہوئی مکو 
رہن رکھا اور ا ےکھوڑ ے سے اک کیو سکیا ایم شن نہیں موی بیہا ں م فک دا بین اور لگا مکوکھوڑے سے ال فک کے من 
کے وا کرد ے؛کیوکلہ زین اور لگا مرگھوڑے کے ماع ہیں اورگھوڑے کے رین میس صراحت کے بغ کی یی وولوں اقل ہو جاتے 
یہ جی بل درخت کے ماع ہہوتے ہیں اور بدو صراحت کیل درشت کے رن میں قل ہوچاتے ہیں اس ل ہک لیم کے 
یے زین اور لگا کا وڈ ے سے ال کک کے رن کے جوا ل ےکنا ضروری سے۔ 


َال وَلايَصح الرَهْنْ بالمَاتاتِ کَالْرَڈائع وَالْکُرًاری وَالمْضَارَبَاتِ ومال الشركة ن الْبْض فی باب 


ید يو رو 


3 5 ا 
پاو و ےر ود ر او 
2 


٥ ۱ 7 2 Ir 9 1‏ ھ2 ۶ 1 رم وو ہے نے 
الرهنِ قبض مضمون فلابڈ من ضمان ثاب ليقع القبض مضمونا ویتحقق إستيفاء الڈینِ منهء وكذلك 
د ہو 


اصح بالَغیان الْمَضْمُوَ ليرڪا لمع فيد ابائ ق الصَمَانَ س بواجب فان د هََك انلم 
: 


دو 


تنجد: فرماۓ ہی سکہ اماناتں جیے وویتیں, عارکیں: مضار بات اور ال کت ےش رن جج نہیں سے وتک رن کے 


7 آنْ اکا جلر(م) UT DIES‏ کچ رین او کروی کے ایا و ال جا 
باب می جوش ہونا ے وہ مون موتا ے ءا ا کا ثابت ہونا ضروری ہے کہ تشون وال ہوجائۓ اور ال سے دی نکیا 
وصولیاپی ہو کے اور ای بی ان اعیا نک رای بش نہیں ے ج وون لر و موں گے دہع ال E‏ ےک ضان 
واج نیس ے چت نھ جب لاک ہدجا ےت بل کی جن کا ضا نی ہوگا ٹس ساط ہوجا ےگا اورشن چک با کا ہے 
"+0" 
اللاتث: ۱ 
الو داع )اا یں طالعواري )4 عاریمت موی رې گں۔ المضاربات ضار بہت کے اموال- 
lh‏ 

ال سے پیل یہ بات آ گی س ےک دک مرن کے عض کم مون ہہوتا سے مکی دجہ ےکم امن کے پاک رمو پلاک 
ہوجاے ذ ا کا قرض سا قط وچا تا ےہ نہیں سے ہہ بات داتع موئ یکی مرہو کون ہونا ضرو رک ہے اورغیرنمضمون سے یش 
راک جا یں ہے ای لیے امام قد ورک و نٹ نے قر مایا امانات یی ورس یں یا میں شار بت اور مال شرت ےش رنج 
یی ے٠‏ کوت رین میں جو ہے ہوتا ے ومون موتا ہے راعش رہ کا مون ہونا ضروری ےتا اک تقض ر مون 
بے درو کی سوا سان ہوجاے :ار چک تین اعا ات موی بوش اس لیے ان ےک 
ر م 

وکذلك الخ ا کا ال ی ےکس طرع خی ممون اشیا کا رہن نہیں ےءاسی طرح وہ چیڑ جوشون ت ہکان 
شون لع د ہو امون ای و ہولڈ اس ےون بھی رن نہیں ے جیسے بک کے قیے می واف ومون ےا نا 
نے کے بد شت زی کے پا کوئی یز رہن رکددی رن چا کک ہے یوین با کے پا ھون اخ ہوٹی ہے کی وج 
ےکا اکر با کے ہے مس جلاک ہوجاے ذ اس پول انیس داجب ہوگا جا ہم ا پا ۰۲ ن 
ساقط وچا ےگا ای ےکی معلوم ہوا کی مون لخر م مون ےاورظا ہر ےک فی رو نک رن یں یں 


ما ايان المَضمُونة بها وهي أن يكو مَضمُوتا بالٰعْلِ أو بالقيمَة عند ملاک مَل الْمَعْصوْب ب وَبَدَل 
مو سی سو ال ا ن الضَمَانَ متقَرر فَإنه إِنْ گان ن انما وَجَبَ 
و وري سے رد وے رڈ ودی ہے 


تَسْلیْمَة ران گان مَالگا تجب قَيمتة قان رھتا بما هو مَضمُو مَضمون فيص . 


زچه: ر ےوہ اعیان ج بذ ات خو رکون ہیں اور ہے س ےکا ی ہلا کت کے ول ا تہ کے یشون ہو کے مخصو بء 
ل امب راور وم رکا فل نت 7 لت ات۴ ہے ؛کیونکہ مان خابت سے چنا اکان ا چ موچور 
ہو ا کی پروی واجب سے اور اکر بلاک موی ہو ا کی ہت واجب موک لپا ہے اہک جن کے کوت رین چوک ومون سے اس 
لیے رن جن ہوگا۔ 


9 آ نال جلر(م) PIX‏ یہی یا رذن اورگروٹی کےا ام مال چا 
مون لعیہ اشیاء کے بد نے ر؟ ن درست ے: 

صورت ستل یہ ےک وہ زم ج ومون غیرد ہوٹی ہیں ان ک ےگ و رین جج نیس لیکن دو چز میں جو مون لحر ول ز اد 
ون میں ان کے کش رہ نک ے او رکون لعی ہکی پان ہے ےک اکر دہ چیزموجود ہو اس کےکی نکی سپ ردکی واجب واو رار وہ 
مود فو ا کی قب ت وجب اکم ہو شا اگ رس یتخس یو و ا و ا ا 
ای کی ی کے ہو لع لیا اور بد لغ لی یکی زی کےکو رک ایا کی نے اپتی بیو یکو بور مکو سا مان دی اورا ی سابان کے 
عون رہن رکا ایا ای ےرا یں کیا او رتال قداص واجب ہوا کی اتل ا رت بر ماگ تک 
لی اوراس پیز کے۶ رہن رکھاگیا فان یش سے مورت شمل رن درست اور چا ے؛کیوککہ بسا ری چ ںون ہیں اوران 
کا ان خابت او رتور سکم ہے چنا اکر م وجو ہو ںگی تو بعیعہ ا نکی روک واجب ے اور امہ ان یس ےکوی جز ہلاک 
` ما ےڈا سکی تمت واجب موی اس لیے اس ہوانے سے باک یز کے تو رین ہوگا ج رون ہوگی اور چون مون ےش 
د ہوتا ہے ای لیے یہا بھی رانک ہوگا۔ ) 
َال وَالرَهنْ ارك باعل لقال ارك جايرة ارق أ الرَهَللاسْْقاء رل ياء قل اوجرب 
وَاِصَاقَةٌ النمْليَ إلى رمان في لتق لا تجوز اما الْك>فَالة ارام المَطالیَةء ر الْتزام الِفعَال 7 
مضا ای الما كما في السُوٰم اء وَلهدا نصح الْگفَالةبعَاَأبَ له على فان راي ارهن 
تر :امھ ی ے ہا رھ ف بای ےک ران پال درک پک ہے اورکفالہ ایدرک چات ے اور( دوٹوں میس )فرق ہے 
ےک رن وصولی ای کے لیے ہوا ہے اور وجب سے پل وول یا ی یں ہو ءاورز ما نکی طر فتملی یکی اضاقت چا نیل ےر ا 
کالہ وو مطالبہ کے التتزام کے لے ہوتا ہے اور ما کی طرف اضاف تک تے ہو کے افیا لکا اتر ا ے جیسے روزہ اورنماز مل ء 
ای لیے اس چک یکفالت جع سے جومکخو ل ہکا فلاں پ تابت ہلان اس کے کت رہن یں ےپ رار شت ری نے وجوب سے 
پیل نی ران پ قتحضہکرلیاادر وہ رم ن شت ری کے پا بلاک وکیا نو امات کے طور پر بلاک ہوگا روتک بی رم یں سے ال لی ےک دہ 
اف وای ہواتھا۔ 
اللغاث: 

م الدرك ‏ پاناءاٹھان فقصان داب 4 پڑے؟آ ے۔ التملیك 4ا کک بنانا۔ 
رن پالدر ک6 عام جواز: 

عل بارت سے پل یہ بات ذ جن شل رس جک درک کے کن ہیں نقصان خسار ہ جن کی کل ہو ےک ای نیس نے 
تی س ےکوی زغ ییک سکن معا لعل اور فا کر نے سے پیل وہ یں و کرنے ا ک ہیں ایا ت مو ای میس میرا نان 


1 ك0 جلر(م) بے رج تی ا اک رن او کرد کےا جا م دسا چا 
ہوجاۓ ونس ای تر دو میں تھا تی رن س7 رکٹرا ہوااورال س کہا ہپ کوک ری سودا یج او راگ رکوئی خسا رو ہوا فو ٹیس 
ا کا ضا ن ہوں ا وکنا پالدرک کچ ہیں اود ہہ چا کر ہے؛ اس کے پا لتق ئل ای صورت مال قل رہن پال درک ہوتا ے اور 
ران پالد دگ جا یں ہے کغالہ بالدرک کے جواز اور رئ پالدرک کے عدم جواز یش فرت ہے ےک جن دی نکی وضصولیا لی کے لیے 
وتا ے اور وجوب سے یلک ری وصولیا یکن ہیں ہے او رورت تل یل چپ معا ل در کگکا ےلو وگ رکیل وچ سے 
ب کو نز واج ہیں ہولی اس لہ شت ری کے ےکی کی چ رک وصوی ا یکن کس ہوکی ء اور ای درک ےآ تر وکل ہونے 
کے اال ےکی رن بالمدر ککو چا ئ نیس قراردرے کے ایک کو زان متا لک طرف و بک درست اد اکل 
ہے ء الل نی ا ھوانے ےبھی رہن پال درک ایی ہے۔ 

ال کے برغلا فکفا کا ستل ےل وکنا لک مقصید ال ام مطالبہ سے اورافعا لکالتز ام ہک طرف و کر سے درست 
ہے سے اگ کوک یفص ز مان مال میں٣‏ 0ھ" در مانے فو ری ےہ ای طرع !کسی نےکصی ےک 
ہآئندہ زمانے می فلاں کے اوی ج تی ترش ےگا یش اس کنل ہوں ت کال ےکک اراس طر عکوئ کسی کے لیے 
رن کن دی رہ کی با تکہتا او رن درس تک ہے ؛کیونکمہ بی دنن پالد دک ے اور رئ پالدرک جا نکیل ے۔ 

فلو قبضہ الخ ا کا ما کی ہہ سک رہن پال رک نے چا یں ےجا اکر شت ری نے رہن رکھا اور جن پال در کا معام 
کرلا عت رھ ع نیں ہواء اس لے گرم ھون شت ری کے پا جلاک ہوجائے ا ای کول ضا نہیں واجب ہرگ کوت عت 
رک ہافل و کی وج سے رامات م وکیا ے اور مانا کا عضا نکس ہو اکرتا۔ 


بخلافِ امن بالدَينِ الموعود وهو أن يول رَعَنَْكَ هدا ِترضَییٰ ال رم وََلَك في کو مه 
حَيْث يك ما سَمّی من الال بمقَابلعةء 7 غ الموعود جعل كالمو جود باغتبار الْحَاكَةء ولاه ای 


وور iP‏ سس وڑھ 


بجھّة وہ و وو ھت حَکمَة كَالمَقبوّض على سوم الضراء فَيْضَمَن 
ترڑچه: برقلا ف اک را کے جوم وگو ری ےو ہواوردہ ےس کہ را من لول کے یں نے ت ٹر ے پال جز ران اک 
و جاک را درہم فرش دیارے اورمن کے قضہ می مرہوان لاک بہوجاۓ تو وہ ای مال کے مو جلاک ہوگا جوم رون کے 
متا سیے می تی نکیا گیا ہہ اس یی ےکہ ب بنا سے ضرو رر موو ومو چو کی ط رع مان لیا گیا ہے اود الس ل کہ برع ہہولن ال رہ نکی 
جہت ےتیل سے جواپنے وجود کے اتبا ر ےکن ہو لیا اسے را کا م دی یا جا ےگا یسے دوسا مان جس پر پھا کر نے کے طور 
نکی گیا ہو پا مرن اکا ضا من ہوگا۔ ' 
سوم سودا۔ طذاقواض رش دیا 

ا ل موو و کوٹ رن جا مڑے: 

صاپ ایر مات ہی نک رن بال درک ہا یں یلین بال وکود کے جو رہن جا ےہ اور اگ ج مال موگور لوتے 


9 اکلہ جلرنم) SRSA‏ رن اور وی کے احا م وال جا 
عقر رن مو جو یں sr‏ م اس ے رورت اور ما چت کے کرت وچ وور ارو ےد ہا ےاوراکر وشت فرش درۓ سے ےی 
ا قر موود کے کو لوگ رن رکھ لے ہیں اور رر د نے ہیں ءا ب اکر کم انس صور تومنو ار دیق تر کا ورواز وبند 
مو ہا ۓگاء اس لیے ضرورت کے تت مال وکود کے جوف رہ یکو چا رازو گیا ہے اب اکر مال وکود ر سے پل رک مجن 
کے پا بلاک ہو جات تو ماس مال کے عو بلاک ہہوگا جم سکیا مرن نے وعد ہکیا تھا راع ٹن بے اتتا بال راہن کے وا ےکر 
لازم اورشروری ہوا > ہوک مال موو دک مال موچورق رار و ےکر یہاں رہ کو چا ارد گی تیا اور ارون موجودہواور گر رن 
مرن کے پا پلاک جو جا ے نو و بین سا قط ہو چاتا ہے اک طرع صو رت ستل می کی مرن نے جس دی نکا وعد کیا تھا دہ دربن 
اس پہ لازم ہو جات ےگا ہکوہ ای کے پا اس دی کا بل تن مرہون بلاک ہو چا ہے٤‏ اور ب مرن نے اس مرون پر ایے ٠‏ 
رشن کے ا ار سے جع کیا تھا جو دی کومو چو ما نکر ہی ع قر ارد گیا تھا ء لپ اس جوانے ےکی مرن بے مال موو وکورا جن کے 
جوا ےکر نا رور ے۔ ' 

صا کاب ا کی مقا ل جیا نکر کے ہو فرماتے ہی تمان ےمان ےڑیک سوداکیا وروی کان 
کے لیے ا ےکر ےآ ی ادراتاق سے و ہگھڑی نھان کے پاس سے فاب موی تا ب نان پا لکی وہ تمت داجب ہوگی جواں 
کوسلمانع نے بنا ٹ یی »کوک 0 پ0 درجردےد ا گیا ےلاک ےم 
ہونے برا سکی تمت بای واجب وی » ای طر ح ورت ستل میں کی مال موو رکومو چووق ر ارد ےکر ل رو رار وا گی 
او چرم یہو نکی پل اکت پم رہن کے ذ سے ا کا برل واج بک ایا ے۔ 


سے ے۔۔ 4 6ھ 2 ص 8 می ي ص دوو .23 ہے عبھ اه 2 25 ۷ مت 
قال وصح الرهن براس مَال السلم وَبئمَنِ الصرفِ والمسلم فيهء وقال زفر تِمژتایۂ لایجوز) لان حکمة 


ڈو وو ہے ہے وور گا ہے ٹھر صر ےر و 3 ددہ در my PI,‏ ۶پ کو رز ان و 
الإستيفاءء هذا استبدًال لِعدم المجَانسّة وباب الإستبدال فيها مُسدودء ولا ان المَجَانسة ثابتة في 


7 
ار ر او د ثر 2 ووو 


المالة فيححقق الإستيفَاء من حَيْث الال وهر المَضموْن على مَا مر . 
ت چه: نے ہی ںک ی سم کے راس المال کے عیب صرف کےشن او رکلم فیہ کے کوش رنج ےہ امام زفر و 
فرماتے ہی ںکہ ا یں ہے ءکیوکہ رہ نکا عم استیفا ء ے اور ہے بدلنا ہے ال لی ےک انت معدوم ہے اوران چیزوں میں استبدا کا 
دروا زس دود ےہ جھارگی وکل ہے ےکہ ابت میں مینست جایت ہے پان جیث المال استیفا ہعطق ہوجا ےکا اور لیت مون 
مول جیا کلذ چکاے۔ 
اللغاث: 

وسلم 4 لک رنھ ی وذروضت [الصرف ہے اند لک ت۔ ظڑالاستیغاء یھ صولیالی_ ظالاستبدال مہ 
بدلنا۔ ال مجانسة چو با م یں ہونا۔ لامسد ود پچ ند 


ات" مم اورصرف میں ری نک 


ضورت مسل یہ کہ ہمارے بیہاں بی سلم کے راس الرال کیش کم فی کے یش او رع صرف کن کک رن 


)0 ابا لر(م) پا ات نے OEE‏ ران او رکروٹی اام وای 

کی ےج بک۔امام زفر بای کے یہاں ان چزوں کے یش رن چائ نیس ہے کیوکہ ری ن اعم استیفا م ہے اور اکر انا چزوں 
عی رمک کو چا قمرااردے وتوا نکی تد کی لاز مآۓ گی تین راس امال فو چ اورمقرر وتا سے اور اس کے کو یھ دوسراد یا 
جار ا ےلب استیفا نت نیس ہوااور جب اسنا نت ق نیس ہوا تو ر کی نویس موک کیرک یہاں است یما ے تق کے مہا ےت کا 

ابدالل لاز مآ تا ہے مگ ہمارکی طرف سے ا کا جاب ہے س ےکہ مہا اگ چٹ کے اتبا ر سے میانست یں ہے تا تم مالیت کے 

اپار سے پات موجود ے اوررن میس وہ مالیت یشون مو ہے اور مالیت کے جوانے سے رن اون صرف اورسسلم فیہ 
وی رہ میس انی موجود ہے اس لیے ان چزوں ےش رن ن بھی ے۔ 

قال وَالرَهنْ بالِْیْٔع باطل لما با اه عَيْر مَمُون تفه قان مَك ذَهَبَ بير شون لا امار 


ےو 


باعل ي قبطا پاذنه. 

تجمد: فرماتے ہی ںک یق کے کش رہن گل ے اس دی لکی وج سے جو ہم یا نکر کے کی زات تور شون یں ہوئیء 
چنانغےاگرمرہون بلاک ہوجاے فو وہ !اخ کی یں کے ہلاگ موی بولگ اف لک اکوئی اتبا رکس ہوتاء لیا مرہون باح کی اجانت 
سے تقبو رہا۔ 


1 | 
e 


ت: 
[المبیع روخ تخد ہ چر۔ طمضمون )ی چ ڑکا ضان دیاجاے۔ و باطل ہچ بے انل ء بے یاد ۔ 

مخ کک رئ درس ت نہیں : 

ال سے بے ہے با تی ےک یشون لخر وکا رن ع تس ہوتا اور بھی چک مون اخ رہ موف ے اس لیے اس کے 
کی رہن کچ نییں ہے ام اکر اس کی با نے مشترکی کے پا کک رکعد یا اود دو رکشت ری کے پاس بلاک وکیا 
شت ری پرکوئی ہمان شلام کی تمت ویر واج بیس موی ؛کیوکہ جب عفد رہن پال وا ت ہوا ےلو اہر ےکا کوک اختبار 
یی ے او رشت زی کے کے ین کی جز ت ده اماٹنٹ کے طور شو ے اور امانات 2 ان ہونے تن ان ان 
واجب ہوا ءا ص ورت ستل یں شت ری لوی صا ن نیس واجب موک 


E‏ ڈووے م 


ےر اد ارحص چدھ عر 9س 0 90 و کیب ور ںا 9.9-2 
وان هَلك الرهن بِثمَنِ الصرَفِ وراس مال السلم في مجلس العَقدِ تم الصرف والسلم فصار المرتھن 


ا 


ر تےو رکو ۔ ہے وس ےرس -“ 7 ےو ر دروا 
موف لین لفق اض حُکُمّاء وإن فرق قل لاك الرّمٍْ بطلا ِرات القبْض حَفيفة رحكمًا. 
نم : اوراگک میکس عقد میں بج صرف کےشن اورک سلم کے راس الال کے کا کن پلاک م وکیا ت صرف اورم تام 
ہوجات فی او دنن کے قراو وصول مر نے دالا ہوچا ت ےگا کوک کا نف ہ وکیا سے او راگ رہن کے ہلاگ ہو نے سے ممل 
دونوں جرا ہو گے و وونوں عقظد اٹل ہوا میں گے اس ےک( تق اورا دونوں رح فوت ہو چکا سے۔ 


7 اك امام Bu‏ جو کب ڈیر AER‏ اورک دی کے ا ضا و سال چا 
إللغاث: 
راس مال السام کے م می ال سباہہ۔ وإ مستوفی پور را یصو لکرنے دالا ۔ و[ تحقق ہت مون ی 
ہونا۔ افعراق چ جداہونا۔ 
,22 کے رک کے ہلاگ و ےکا ان : 
صورت متلہ ی ےک ہاگ رق صرف می کک کے بد رین رکا گیا بات ٥لم‏ میس راس اکرال کے عون رن رکھا گیا اور تھا شک بین 
کیک بد لے سے پیل می شی مرمون بلاک موی نوج صرف اورل گل ہوچا یں کی اور نان اپنے دی یکو وسو لک نے والا غار 
وگ مم من کے تقد می لاک ہوکئی سے ای س کہا پمرٹ نکاعکم ف ہو کا ہے ادر تن سے تنعل مو ہا سے 
اس لے بے بھ یگل ہوگی اورم ٹن ا سے دی نیکووصو کر نے وال کی شا رکیا چاسے گا ایت اکرش مرہون کے بلاک ہہونے سے پیل 
ھی راک اورمنجن دونوں جداہوگنےتذ وولو ں بیع ال ہو جا می کی کیرک اورراس امال ےر تر تیت م ہوا ے اور نہ بی ما اور 
رون تخ ملاتا ہہوئی اس لے ای سورت میں وونوں کے پل ہوا کی ۔ 


رر 
9 یھو رر ردھ و گ ہےر رر ووي و رو سے د ےدے 


وان هَلَكَ الرَهْن بالْمُسلم فيهء بل السَلَّم بھل کہ معنا أنه ضير موف لِلمُنلم فيه فلم يى النَلم 
ھا : او راکم زی ےک دالا رک بلاک ہوا ےآ ای کے بلاک ہو نے سے کی کم اکل ہوجافۓےککی اور ایکا مطلب 
ےس ےک ردب اسم مسلم فیکووصو لکر نے والا مہا ۓگاءلیذاعحقیسلم باقی نیس ر ےک ۔ 
مربروضاحت: 

مورت مل یی س ےک اکر دولوگوں نے آ بی می تس مک معامہکیااورعتناۓ عق کے مطا بی مال ن می سے ایک نے 
راس ا مال دوسرے کے جوا کروی اورا نے سم فی کے جو راس المال وائے کے پاس اناو کی سا مان دن رکعد ا و ہے 
صورت ھا ہے اب اکر دہ سا مان جوسلم فیہ کے موس رن رکا گیا تھا تن کے پاش بلاک ہو ہا سے تو عق کم اٹل ہو جات گا 
ادرا کے پل ہو ےکا مطلب بی ےک عق سم ہام اورگل ہوکش وکیا اس لیے رب اسلم نے سم فی کےےکوش ب نکیا 
اورووال کے پاک بلاک ہ وکیا تو اہر ےاس برا سک کی ت ہدیا سے اوردہ ای ےو حکووضصو کر نے والا وکیا ے اس لیے عقر 
متام ہو جا ےگا۔ 
ولو تَقّاسَعًا الِسّلَمَ وَبالمُسْلم لہ رهن يون ذلك رتا بواس الْعَال ختی يبء لته بَدَلَُ فَضَار 
امغوب إا َك و رَه بكرن ره نج . 
چه: وار عات ےی مور کردا اورسلم فی کےموس رن تھا او وہ راس الرالی کے۶ رن جو جات ےگا بہاں کک 
کی ک7 ہو ن لوبو کر لگا ء اس لی ےک راس الما کم فیک برل سے نا الما ہوگیا یی مفصو ب جب ہلاگ ہو جا ۓے 
اور ای کے ویش یسر من مونو وہ ا یکی شمت کے کش دربن ہوگا۔ ۱ 


0 ااا KR PR O‏ او کروی کے اظکام و سال ٤:‏ 
اللَات: 
ل[ تفاسخا) بات د ےا کردیا۔ المغصوب صب شدہمال۔ وات خیس روکتا۔ 

م کے ہو ےکیاصورت یں : 

۱ سورت ستل یہ ےک اکر ور رت مسل وت ہو جو ما کی ا یہ ےک کن ہواور عا مین بل رکوس کر وی9 
وو رشن تو لم فی ک ےی تھا وہ راس ال یال کے کش رن ہو جا ےگا اور رب ام کو بین موک کہ جب کک را ئن اک رای امال 
ہد ےا کی وف کک وہ اک کے کو سن م رمو نکو ا پنے پا کی ردک ہے یوت رای الال یکا ہدل ےاوررب م م زر 
رو ےکا تھا 0 ,0+0 ا ۳ھ را 
مفصوب منہ کے باک مفصوب ےکو لکوئی رن کہ دقو ہے جا سے اب ارا صب جرا ہے اس کے با یی خصو ب بلاک 
ا ےووہ ران جو ممصو ب کش تھا اب بد ل کر ای کی تست کے وش رن ہو جات ۓگ کوت تت بی مخصو بک برل ے٭ 
اک ط رح سورت ستل می بھی جب سلم فیہبلاک ہوجائے تو راس الما چون ا کاپد ہے اس لیے ای ےو رک ہوگا۔ 


وو ا 


7 رو 2 71 دو وي ,و ر کرو 0ن وس رر و ہیں کی پل کے 
ولو هَلَكَ الرَهُنْ بعد التقاسخ يهك بالطْقام الْمُسلم فيه نه رَه به وَاِنْ گان مَحبوسا بعر كَمَنْ بَاع 


َا وَسَتَم الع رحد امن رَه ف تَا ال أن بَخبۂ لذ ابيع ن القن له وؤ هَلَكَ 
الْمرْهُوْنُ بلك بِالكمَن لما ناء وَگذا آو اشْترٰی عَبْذًا ِرات ادا واڈی تَمَنَه لَه انْ يَحْبِسّة لیستوفی 


رو ےر سے 


ال َء م َو هَلَك الْمُشتراى في يد المشتري ي يَهَلكَ بقيمته. 
نت :اور اکر عق ریلم کے ہونے کے بحرم رمو ہلاک ہو اس غلہ ک ےگ بلاک ہوگا جو سلم خی ہے اس سل ےک یرای کے ۱ 
یٹس مرہوان ےا E E E‏ و شس نے لام یی اور کو سیر بر کین کش رین ن ےکا 
بر عافد بن نے تع اتا لک ر لہا باک بن کہ وو لے کے لیے مہو ورو کے ر کے اس لی ےکن ا یکا ول ےء او راگ 
مون جلاک ہو جاۓے نون کے کش بلاک ہوک ا وم یکی وج سے جوم جیا نک کے ہیں۔ 
اورا لیے بی اگ ری نے شرا فاسد کے طور بر تلام خر بوا اور ا کاشن ادا ءکردیا تو شت ر ی کون ےکن بصو لک ر ےکی 
خرس سے کور کے ر کے پچ اگرخر یرک ہوئی چڑ شت ری کے پا ہلاک ہوا ے ڈو اپنی تمت کچ ہلاگ موی _ 
اللات: ْ 
التفاسخ 4 کرا۔ تقایل با اکر واف مکرن 7 20ء" 
ےپ یآ نان 
مورت متلہ یہ ےک اکر عاق بن کے بی سمل کو کر نے کے بحدمرہون لاک ہوجاتے فو ماس طعام کے بد سے ہلاگ 


9 ابا جلر(م) بل رم BEER‏ رکردیی کے ا حا ورس انل جا 
ہوگ جود رت قیقت سلم فیہ سے اور اصلا مرمون ای کےکوٹش رن ےگ چوک کے بحم رہون راس الال کے کش ران موی ای 
یے بے وتم وکنا تھا کمرہو نکی ہل اکت راس امال کے کون ہ ومن صاح پ کاب نے یھلك بالطعام المسلم فی ہک ےکر ال 
وم کور ار اور تروک دیا اورم ہو نکی بک کو صلی عرض من سام ورک طرف شو بکردیا۔ 

صاح پب کا ب ا کی ایک شال یا نکرتے ہوت ےرات ہی کشا سلمان نے نھان کے پات ایک خلام روش کیا اور 
فلا مکوشتری ق نمیا کے وا ےکر واکان ج بن لی کی بار کی نو مشتربی ن ےشن ےش باک ی سلمان کے پا کو 
رن کر دی »ای کے بحدسلممان اورنممان نے اتاق راء سے ۶2 کرویا نوع" یی سلما نکو بین ےک ج ب کک ابناخلام جو 
سے اسے وول ہک نے اور شت زی سے وائینل نہ نے نے اس وق کل ا یکی ر یا من کی و چ 0 
٠ن‏ کا برل سے اور تی کا اقا رک لی ےکی وج سے چون نک مطال یکر معدوم ہو کا ہے اس لیے باع ٹن کے برل سی یی کی 
ریا کے لشت ر یکی رن ری ہوئی چ کاپ پا روکے رک کا دا ہیا *اوراگرمرہون با کے پا پلاک ہو جائے تو 
ا ک ہلان ےک ہوکی او راک رن ہول ےکی وجہ سے مرو نک کے بد کے کو ھا ہم اس کا اص لج نشین ہی کے 
یس تھا اس لے ا یکی جلاک ی کا متنا کل صن بی ہوگا ای ط رح صورت متلہ می بھی اکر چرم رہون راس امال کے توش کو ت مر 
ا کا مس ای جوک لم فیہ ےو نھااس لیے ا سکی بلاک کی لم فی قی کےے کی شار ہا ےک کت 

وکذا لواشتریٰ الخ ا کا اکل بے جک اگ ری نے شرا سے فا سد کےطود پش کی خلا خر یر اغلام بر کر کے 
ا کا بھی ادا ءکردیاال کے بعد عاق بن نے ای ئ کور کر جا اق شر یکو یقن ےک ج بک بال سے وہ انان وصول 
جن فک لو کر سرت ےھ مض ون کر ےاورا کان 
دی نکی طرع ہے لپذا شس طرح مین اپنادین لے سے پیل مہو کور کی کات رکتنا ہے ای طرح صورت ستل میں شت ری کی 
انان ین سے پیل فلا مشت رب یکو رو کے رک اع دار ہوک اور گر وہ لاھم شت ری کے پا ہلک ہہوتا ےا دہ انی ہت کے جن 
بلاک موا پا شر یکو چا ےکہ پل وہ غلا مکی تت اداءکرے پھر با سے انان وسو کر ے_ 

وا ر ےکی یبھی چک جو بازاری بھا رتا ہے اسے تمت کچ ہیں اد ا اور زی می جم ےکرتے ہیں اسے 
تی نکھاجاتا ي 


ال ولا يجوز رهن الجر والمدير رَالمُگاتب وا لی لان حَکُم الرَّهُن وت يد الامتیقاء وَلابتحفق 
الاستيفًاء من هو لاء لعَدم الْمَاليَة فی الْحَر وَقیام المَانع في الَْاقينَ . 
تھا : فرباتے ہی ںکہآزادہ یدب مکاحب اور ام ولدکورن رکتا چا یں سے کی وک راہ کا یر اتا کاشموت ہے اوران 
اوگوں ے ایی ن یں ہوک کوک یس مالیت معدوم ے اور ہا س باح مو جود ے۔ 

اللغات: 


ارآ زادشریف۔ ادر وہ لام ےآ تا کی موت کے بعر زاد ی ہو۔ الم مکاتب 4 وہ فلام ے 


7 آنْا بے BERA SSE‏ رین اورک ر دی کے اکا و ال جا 
ال ےش زادی کی ہی شک یگئی ہو جڈام ولد ۱وہ نکی نس ےآ تا کی اولاد بیدا ہوجائے۔ 
آزادمیر:ءکا جب اورام ول دکا ران درس تکڑل : 

صورت مل یی ےک ازاھ او اتب وین نای ہے یکی تیا هد بوت سے اور بد بے 
27 کا یں ہے ا لی ےکآ اد شتو مالیت کی کدی سے اور مد پر ویره میس | ا 
ین دجن تر یت راقی سای لے ان سے استیا کان شل ؛لپذاان ےئش رین رک کی وسیل سے ۔ 


ر۶ودھ رچدھ 


و يجوز الرهن ب بالگفالّة ية بالنقُس وکا بالْقَصَاص ف في الف وماد وها عر اإسييايء بخلافِ ما دا 


رو دو SI,‏ ٹر وت ےب دوے 


گان الْجتَاية خط ن ياء ارش من ارهن ممن وَلَايَجُور ارهن بالشفعة لن المع عير مَضمَوْن 
لی المشتّري وَلَ‌اَبد الاي وَالعيد ديؤن مدنت عر مون على الولىء انه لو مَلَكَ 


و ر سد dos‏ 


لامجب عليه سىء ولا باجرة التائحة وَالمَیيَة تی لو صا ع لم نممو نه يقابل خی مَضمون. 
رزچه: اورکغاات پاش کے عو رن دکنا چائزنیشل سے اور ایے بیس اور مادون انس کے تماش کے می رہ جائز 
یں ہہ برخلاف ا صورت کے جب چٹاییت طا ہو > یرتک لن سے اش کی وصولیا کن سے اور شق کے موس ران رکھنا چا کر 
نھیں کتک شت ری پر نیرون ہے اورعیر انی ادرعبد ماذون اود مد لون کٹ رن رکنا ا ہیں ہے یوک ہیموی بر 
مضمو نیس ہوتا چنا می گر ہے ہلاگ ہو جا ے موی بر نیل واجب ہوک اور ئ تی رو کے اورگا نے وا ی گور تکی ارت کے عیفش 
رصن چا ےک گرم ہون ضا ہوجاے قد فمو نکی ہوگا ال ےو یی ضمون ای کے ما یں ے۔ 
اللغاتث: 


تعر پ نل ہوناء رشوار ہو ۔ فڑالعبد الجانی چ جناحی تک نے دالا غاا م اجر ة النائحة نو ےکر نے وا یی 
ارت ولا مخخیة گا نے وای _ 
کفاات )شض اورقا س میں رین درس : 

صورت مس نے سے پل ےکزالہ پان کو ہے کفالہ پاش ہے ےک گر یتخس ےکوی مقرم و اور اس مقر ے میں وہ 
راد ہو اورا کی کے پھامگ کا خرش وین دوسا دی ىہ کی ےک بی اس کے نہ با کی گا ری لیت ہوں اک وکنا ر اض کے ہیں 
ادر ای سمش رن رکھنا چا ہیں سے ای طرح قا پات مین ترآ اک یکو کرنے سے تال پر جوقصائس واجب موتا ہے 
اس عا ۶ں ےک بھی رن رکنا ہا زلیس ہے اک طرح قداص پاش ےکم جم خلا یھ ےج رکا ات کاٹ ویاو زی قح رکا 
تما داجب سے اب ال قمائص ےک رن رکھنا ہا کہ کد سے :کوت رہ کا م ید استیڈا شی ہش وصولیاپ یکا جوت ے اور 
فصا ی ے استینا ا ےا 

اس کے برقلا ف اگ کی سے کی سے دوسر ےکا پت ھکاٹ دیا چان سے مارد اورا یکی وج سے ہرم ےر دیت پاش ن 


ےہ یت 
ہے اس لیے اس ک ےجو رک رکھنا درست ے۔ 

ولایجرز الخ رات کشت ےش را ہنا چی وی ہیک نامز پر یں مون اٹاک ری 
شس نے الک ز مین فروخت کی جودد یا کےکنارے ہواو رض کے شف طل بک ر نے بشت ری نے اس اویل مشفو ےہ کے وف رک ری 
ارح ن سے »یوت رہن مول نے ہوا ے اور مون چڑکا 31 ہوتا سے اورصو رر ستل ہیں شت زی براس ارس مشفو کاضان 
یں وخب سے جا نے خر رذ ہے+اس لے اس و رہن کی یں یپ 

ایطرب! سی موی کے فام دا اگ داجب ہواوردہخلام سی مکی اوش میں موب ہو موٹی کے لیے اس کش ران 
رکنا درست اور چا یں ہے ؛کیونک رن ضمون رکا درست ہے اور رفلام عو کی ہےء چنا اک ہے لاک ہوجائے فو سی کے 
موی کول ضا نیس واجب ہوگاء لپا جب خودفلامنلمو یں ہن چلراس کے کوش رہن تھ یسون جن کیو ںکر درست ہگ ؟ 

ای طرح مقر فلام س ےم بھی رہن رکا یں ہے ؛کیونکعد مقر و بھی نمو یں ہوتا اور ہی ال سے دی نکی 
وخولی انی مون ے۔ 

ولابأجرة الخ اکا کل یکذ یھ ےکی میت پردونے والی کور تکوکرانے پرلیا ای شاوی کے موتح گے 
وا ی وراو کو بلا اورا نکی ا جرت کے ۶ں ان کے پا کون چ ز جن رکودکی یرک کی درست اور ہار یں انت ان 
وراو ںکواجرت وک ی ںی تو پچھ راس کے متقا بے می سکوگی ادفی ہی چیزنییس موق چہ جات ےک ای کے مقا لے میں رک یں 
شون چچز ھی جاے ء نی وجہ ےکا نکی ارت کے مقا بے یں اگ ان کے پا کو زین رکددیگئی ادرو ان کے قیضے میں 
پاک وی فو ال پر رن کے احکام ہار یں ہوں گے اور ای لاک تک وج ےا نگورتڑں باو صان واج ب کیل ہوگا- 
ولا جوز یم أن يرهن مرا أو َرَعتَة مِنْ سم و می 2 اإإْقَاءِ وَالاسْیيْقَاءِ فیَحَت نلم 
الراهن ! اا گان ذا فَالحَمر مع مَضمون عليه لذي كُمَا ! اذا غعَصبَةُء وان گان ارهن دمي لم يَضمَنهًا 


ٹر ووو 


لیم گا صتا قصب بن بف مالا جری ذلك و بهم نا ال في عم ____ 
تر چہ: اورمسلران کے لیے دو شرا بک رک رکھنا ہا تد سے اور نہب یکی مسلمان یا زی سے شرا بکورجن لیا پاک سے کوک 
ملمان کے میں شرا بکود ییا اور لینا حع ر ے پچ راگ ررا جن وی ہو ی کے لدان پی شراب مون موی بے اا ی صورت 
س جب امان نے ف یکی شراب نحص بکی ہواو رار مرن ذمی موتو وو لمان کے شرا ب کا ضا کک ہہوگا کے ای سورت 
ضا یں ہوک جب اس نے سلما نکی شرا بحص بک ہو۔ 
برقلا ف اک صورت کے جب عق ؤمیوں کے ما ان جا ری ہو یوت ان ےکن ہیں شراب ال ے۔ 

شرا بکا رن یناد یناور ست : 

ص وریت ستل یہ ےکرمسلمان کے لے دت شرا بکورئن د ینا ہا ے اور تہ یکی مسلمان اور ذئی سے شرا بکورتن لین 


1 اپا جررم) 5 سک SSE‏ کی یہ 7 کک دک اورکردی کےا ام وای ۲ 
جا ا سے یرتک کت رن اور جواز رہ کے لیے لین دی ن ضرو ری سے اورملمان ےکن یس شراب کان دم نوع او تع ہے۔ 

ٹم الر اهن الخ ا کا ماگل ہے ےک گر ذئی اور امان کے درمیا ن قر برعت ر رک منعقد ہوا اور ی ممسلمان کے پا 
ررکن رکھا اور وہ لمان کے پاس بلاک موی تو مسلمان اکا مان کل تمت داجب ہوک ءکیوکلہ ذمیوں ےکن خر مال 
ہے جی اگ رکو سادا نمی و یکی شرا ب فص بکر ےت اس کی تمان داجب ہوتا ت 

ا کے برخلاف اکر ران لمان ہو اور اس ےکی ذگی کے پا ر رن ہو اور وو شر اس ذکی کے پال لاك 
ہوجاۓ تو زی پا ن یں واجب ہوگا کیو ملمانٰ ےکن میں نھر مال یں سے می وجہ ےک اگ رکوئی و یی ملما نکی 
شرا ب فص بک لے تو اس کی عضا ن یں واجب ہوتاء ہا اکر دو میوں کے درمیا ن شراب پر رہ یکا معا ہوا درست اور چان 
سے اور بلاک ٹکی صورت شون نع رخان واجب ہوگا یوگ رذمیوں ےک میس مال ے اور چب ہے بال ےلو ظاہر ےکلہ 
مون “ی ہوگا_ ۱ 


7 2 
2ے وہ بمو ے 5 7 سر و یتہر E‏ اا 9و9 CEE‏ در 2و و 
5 


ئا يقست بال عِندَهُم قور رنه ورانا ما بم گا جور فيم ن لسن 
:رہام دارو دہ ذمیوں کے یہا ںبھی ا یں ےہ ای لیے ان کے مای کی مروا رکو لین اورد بنا جا زی سے جیی اک 
مسلمانوں کے درمیان جائ یں ہے 
مروا رکا رم نی کے بھی ورس یں : 

ستل یہ ےک شراب تو ذمیوں کے بیہال مال ہے اس لیے اس دان رکا ان کے ییہاں جا ہے مان ینگ رم رداران کے 
یہا ںبھی مالینئیس لزا جیے جما سے بیہاں مردارکو رہن لیا ینا چائزنیل ہے ای بی ذمیوں کے بیہا بھی مردا رکون ینا دا 
بال ہے۔ ۱ 

ثر دو وخ 


ر کے کرک سر گ دووں ۶ ۶ی کا سر سیر ر 9ر r‏ ت روہ“ 
ولو اشتراى بدا وَرَحَنَ بعمنه بدا او خلا أو شاة مَذبوحة ثم ظهر العبد حرا وَالخُل خمرا وَالشاة ميتة 


4 2 3 5 سے ےک .5 2 ا یس ے5 نے ہے سے سے 3 9 72 
ت م 27 ت 

ہے و ص 4 ساب سے سریۓ >٦“‏ ےج سر ىر ہے می پررپ ایی ا ىر ر اکا ا ر ر 4 
وَھٰذَا كله على ظاهر الرُوَایّةہ وَكذَا ادا صَالحَ عَلی إنگار وَرَهَنَ بِمَّا صَالَحَ عَليه رهت م تادا أن لين 

صرح سب ۳1 م ۰ 
9 3 مووي رر در اھ e‏ ر کت د_ ي و 3 
٭ے ٠‏ سے 2 7 7 7 5 ٠‏ 7 .۰ 
لن جم : ورای نے ملا خر بدا اراس کے کے کوٹ خلا ء یا مرک یاذ کرد ہ جک ری وحن رود یا پچ ملا مآ اد لاء رکم 
ا اور ری مر وار قو راون موک یگ شت ری نے اپےے رہ کے بد لے دن رکھا تھا جو اہرآ واجب ہے اورا ہے بی جب 
کی خلا مکو کر کے ا کی تمت ک ےجنس رن رکھا یمرو غلا مآ زا لکلا اور بسار بجت ظا اروا کے مطا بی ے۔ 


اورایے نی جب انار کوٹ مرا لم کی اور یز رصاح کی اس کے وٹ رہن رک دیا بجر وولو نے قرش کے تہ 


1 آ ال جلر(۴) 7۲ ESE‏ کت کے اوک کے اکا وس ائل جا 
ہونے باتفا قکرلما تو بھی رہ مون ہوک اورتضرت امام اید لوف لی سے اس کے خلاف مرک ہے اور الیے بی ا گنس کے 
پیل مسائل می بھی ا کی تیا ی ہے۔ 
اللغاتث: 

الل ر وشا ری فانصا دق 4 بام کی با تکی تحمد ا نکن :ن ہون_ 
اگ رم رمون غلا رآ زاوخایت موگیا ت کیا 
ال سے پیل ان ورتوک بیان تھا جب مرہو ن کا پیل کی سے7 ی ر می ہون معلوم ہو نان اکر لے سے می با س نہ 
معلوم ہوں اور یش نے لام شر ی رک اہی کین کے نلام یا کہ اذ کرد و تر یکو رہن درکھا اور بعد بیس اہ رہ اک عبر 
مرون آذ اد ے یا رک رمو شراب سے با شا م رمو میید اورمردار ےل ان تام صورلں ن کون اء بان جن 
سے برای کو اییے د ہیں کے متا بے میس رک رکھا گیا تھا جو ظا ہرد باہراود واججب تھا ای لیے رکون جہوگا اور ہلاگ ہو ےکی 
صورت ں فلام کے اور عبد مرمو نکی قبت می جو چیک مالی کی ہو دہ واجب موی ۔ 

و کذا الخ الک اکل ہہ ےک اگ رین نے لاکوی خلا ما لکردیااورا کی تمت ےکوی چ رئن رکددی کر 
بعد میس ہہ بات سا نآ یک متتو ل ملا میں 0+“ 0 پیک رن ن کک کی کے وقت رمو لرن 
وای کے بد نے رن رکھا میا خھاء اس لیے رہن کون ہوا 

ای رع اگرفتمان نے امان پر دس رو ےکا وکو کیا اورسامان نے پیل اکا رکی اکر ج باو و یس میں ہو ےکی تو لہاان 
ن کہ دیک کیک س ہا د سے دک دو پے می رے پاس ہیں اس کے عی ایم رمصیا لس کرو اور اس رہن رکرلوء اس کے بعد 
وولوں نے انفاقی رائۓ سے ہے ےک رمیا کہ سلمان تمان ٤‏ کون رض یں تھا تو بھی رن مون ہوگااو اک تلم مون بلاک 
ہوجاتئے و من پر ا کا تان واجب ہوگا ہکیونمہ بوقت رہن و وکن وا نی کےئوٹش رن رکھامکیاتھا۔ 

صاپ برای ےرا کے ہی کہ ورتا متیر ت اہر اروا اور ور عاي , سل ونب طا ہیں ورت ہآ ری 
ستل یش امام ابو لوسف ول کا اختلاف ہے چنا چ دوفرماتے می ںک جب راک اور مجن نے عدم دبین اشا نک لیا و ظاہر ےک 
ا نکیا اشاق عدم ضمان می ںچھی مو وکا اورم ہو نمضممو نکہیں ہوگاء انس کے میس امام ابو وسف لٹ کے اتا کا تقاض بے ےک 
انل کے تنوں ستلوں می ںبھی ا کا ہی اشتاف ہو 


ر 2 گا و لے ا مھ ےڈ 5 201 ر ۰ ا 3 و ١د‏ سر س ن 
قال ویجوڑ للاب ان يَرَمَنَ بدين عليه عبدارلإبنه الصغير لان يمك الإيداع» وَهٰذًا أنظر في حَقِ الصبي 

4f‏ ت ص EL‏ سر سے سے .- اس ت 2 روت E‏ ب 
مهن فام ارهن بجفظه آَم ية العرامَةء ولو عَلَكَ يهَلَّك مَضمُوْن رَالرِيعَة هلك أمَانةء وَاْرٍّي 


7 ہہ 3 ا و ےچ - اک ر یر 3 £ 2 ود الہ کک اڈ سرع دھ وس ڈو گی ہین 
بمنزلة الاب في هذا الباب لما بيناء وعن ابي يوسف ية وزفر يليه انه لاإيجوز ذلك منهما وهو 


2 3 کرت وی او و ھا امو س١ا‏ 4 ا ا EE‏ 5 فور مہ وت و6 2 وم رت 
القیاس اعتبارا بحقيقة الإيفاءء ووجه الفرق على ظاهر الرواية وهو الإستحسان ان في حقيقة الإيفاء اِزَالة 


) 022 جلر(٣)‏ 2 ھک رھب ت۹ 7 رن اورک وگی کے اجام وال ( 


ڈوو 


ملك الصغير من غير عرض يقابل في الالء رفي هدا صب حافظ ماله نََجرًا مَع بقاءٍ مله فوضح المَرْق ‏ 
جات رر ات ج ےت تی ھت تہ 
رک ےکا مالک ہے اوررئن دکھنا پچ ےن ٹس ایداغ سے زیادہباع شفقت ہے کیوکہ وان کے وف سے ع تن ای طرح 
مہو نکی تفاظ تک ےگاء اور ار جلاک موا تو مون ب نکر پلاک ہوگا ج بک ود عت اماخت ‏ نک ہلاگ موی اور اس باب یل 
وی باپ کے در ہچ ٹیل سے اس دم لکی وج سے جوم جیا نکر کے ہیں ۔ 
ضرت امام ابو لوس 25 وش اورامام زفر بھی سے ردک س کہ باپ اور ی کی طرف سے رک رکھنا ان 
ایفا کا اتارک تے ہو سے قا بھی بی ہے۔ ۱ 
او راہ ر اروا ہے کے مطابقی وجذرقی ہے ہے( بی اخقسا نبھی ے )متا .2 ں کے لیر صصق کی مکی ت کا 
ازال ے چون الال اس ملک کے مقائل ہو اور ران رک بیس ا یکی کی تک بقاء کے ساتحعد سا فی فور اس کے مال کے لے 
7ر فو ےرت 
اللغاث: 
الایدا ع ابات دکھوانا۔ طانظر زره فقت _ لإحيفة الغرامة ٣وا‏ ن کا ان يث 
کے کے ال کر کنا : 
صورت ئل یہ کہ باپ جس رح ای یر ج کیا جا کا ول او رر رست ہونا ہے ایر اس کے مال اور ویر 
80 ۶و سرن کک ر 
وداج اوراخیار یکی ہے ےی ا اکرصنی کے ما لکا کا پاپ رک د کے ذ کی جائز سے اور صرف ہا یں پر وداعت 
سے نل او ربت ھی ہے اس ل ہک ود لت کے بالتقائل رہن میس ےکا مال زیادہحفوظ ر تا ےکی وک اکر مال ہلاگ ہو ہا ےو 
مرن پا کا مان اجب ہوتا ہے؛ ج بک ود اعت ٹس بلاضان مال لاک موتا ے نیم نون ہلا ات کے خوف ہے مان کے سجب 
ایی رع مال مرہو نکی اظ تکرتا ے ج بک مودغ مان ےکن رجا ے ال لیے یاد نوجس د اء لپا اس صورت میس 
نر شفققت زیادہ ےہ اس لے اس جوانے سے رجن ددیعت سے ال اور برت سے اور طرح پاپ کے لیم یر کے مال 
کو رہن رک جا اییے بی وی کے لی بھی ران رکنا ہا تا ے »وتک اس لیل میس وی باپ کے تام متام سے اور پھر دہ 
وی رھک الک ے زار ا و اوی ما کک موا _ 
وعن ابی یوسف الخ ا یکا اکل ہے ےکہامام ابو لوست وای اور امام زفر ہیی کے بیہاں باپ اود وی دغیرہ کے لیے 
نر کے ما کو رئ رکھنا ہا نکی ہے اور تیا بھی ای کا متا شی ہے دجہقیاس ہے س ےک جب باپ وغیرہ کے سر کے ال 
سے اپنا فرظ ادا رک رنا ہا کل ہے نے رہن درکھنا کیے جات موا ے ج بک رن می لبھی می بات سے اود ووی ایک طرح ہے 
قر ضیدجی اداءکرنا ے۔ 


9 ۽ ناما بر 5ی .یتہر راکرد کے اکا 2 

ووجہ الفرق الخ صاح پکتاب تیا ی مم اورنظا ہرالردایوا تان مل فر کے مو کے فرماتے ہی ںک با قر ادام 
کو لوزن 7ر وت ہے اور تی رولو ںکوای ک ما درست ے؛ بل وولوں میں فری ےاوروہ س ےک تر ضارا 
کر نے ٹیل مخ رکا مال بلاعیش اورمفت زال موتا ے جج بک من رک میس د بن بای عون کے بد نے دیا جا تا سے سا تد ھی اتر 
ران یش اس کے ما لکی حفاظت میا مت کے لیے ایکگگراں او مہا ن کی مقر رکیا چا ےہ اس لیے اس جوانے ےق رض ادام 
کرنے اور ری رگ یں فرقی ہے اور وولو وای امتا فط ےء ای لیے م کے ہی ں کسر کے مال سےقرضہادا مکرنا ار یں 
یں ےت م اسے رک رکھنا درست اور چا کے - 


رادا جار الرَهُن يَصير ارهن مُستوْفَ ديه لو لَك في َہ+ وَيَصِير اب أو الرصي موف ل يضم 
للصبيء اه قعلی دی بماله وَگذا َو سَلَطا المْرْتَهنَ على بیٔعہ جو بی و بک ف 


و ا و ا 


الْمَسْنَالَة ة الع فان الأب 1 الْوْصِي ادا باع مال الصبِي مِنْ عَریٔم فيه جار رقع لْمقاصة 


وَيَضم يضمَنة لبي عِندَهُمَاء عند ند بي عَبْقَة اي لا تفم المُقَصَةٌ رگا وکیل الع بالیٔع ء والرهن 
نظیر الع ترا الى عَاقیته من حَيْثٌ وجب الضمَان. 
ترتج: : اور جب رہن چا ےن اگ رم ہون مرٹجن کے قت میں ہلاگ ہو جائے و ھن اپنے دی نکوصو کر نے وا ہوا ت ےگا 

اپ کن = E E E‏ ان 
ال سے کے بال سے اپنا قر ضر ادا کیا وی اا و ر ا 
کی2 NE‏ لک یں۔ 

حقرات مشار فرماتے ہی ںک ا س مت کی ال کی ے ہے چنا نچ باپ بای اکر ےکا مال اپنے ترش خواہ کے تفر وت 
کروی نے چان ے اور مقاصہ وا ہوجا ےگ اور رات طرف ےتا سے ا ا ا لے سےا 
ضا ہوں ےکن امام ابد لیسف وخی کے بیہاں متقاص نیس وا ہو e‏ ل 
قر ے وجب مان کے جوانے سے اس کے اما کی رفظ کر ے ہو 
اللغاث: 
پمستوفی چ وصو لک نے والا ۔ فمو فی چ لرا نے والاء اواس یکر نے والا۔ لإغر یم رش خا المقاصة) 
برای سراپر اوا یکر د ینا 
ےکارکھا ہوا رک پلاک ہو جا تو ا کم 

یبارت ال سے م ربوط ہے اور ا کا حاصل ہی س کہ جب تارات رشن با سے یہاں باپ اود دی کے لیے چے 
کے ما وران رکھنا ہا ہت اہر کرای مال پک کے اکا مکی جار جہوں کے چنا مہا اکر وہ مال رہن کے ت میس ہلاک 


چا 


0 02 جلرزم) 1 مر GALE JE‏ ® و رشن اورکردگی کے اکا دای چا 
ہوجاے مرن ا دی نکووصصو ل کے والا و جال ۓگا اور باپ اوی دونوں میں ے جورانن موگا وہ د سے برک اوراے ادام ۱ 
کرنے والا ہو جات گا گر چک یق رض مر کے مال سے ادا ءک یا گیا ہے اس لیے ادا کے وانے پر چے کے لیے انس کے بال 
کاضان واجب ہوک راہ وہ پاپ ہو یاڑٗی- 

و کذا الخ ا کا ماگل ہے ےکہ باپ اور یی کے یمن کے ما لکو ی کان ہے لبذر اکر وہ دولوں پان یش ےلو 
ایک مل غر کے الا ر صا کرد ےل یک درست اور چا ر ENIS‏ ے اور باپ اوروی 
رولوں اس کے ما کک ہیں :اس لیے اا نکی طرف سے او وکیل اورسلریا درست ے۔ 

قالوا الخ رات مشار فماتے ہیں کرات ط رشن چا او امام ابد برست لی کا ےاخلاف ورال ب کااخلاف 
ہے اورا کور بھی جوڑ دیاگیا ہے تین بش ان را تک اختلاف ہے ےک اہ پاپ یا یھی دوفوں یش سے کی پر دوسر ےکا 
شرضہ ہواور پچھ رم روش فرش خواہ سے نر کے ما لکوفر وخ ت کر ے نو فرش خواہ مج نے ےکا تا ےت بش نک ماص 
ہوجا ےک تن رش کےا ون یٹ ہا ےگا 

اس کے برخلاف امام اب ولوف ولٹ یڈ کے بیہاں کے تہ ہا تد موی کان مقا صت ہوگا بشت ری پیش کان داجب ہوگا اور 
ا سک قرضہ بدستور ہا رےگاء ایی ی اکر زیلدنے بکرکو اپ اکوئی سا مان فروش کر ےکا وکیل بتایااوربکر نے تیان کے پاک سے وہ 
سامان تی دی اوربکر تجا نک رض تھا تو حرا ت ط رشان چا کے یہاں مقاصہ ہوگا اورنھمان پش نکیل واجب ہوگا ج بک اام 
اب ولوف وی کے یہاں متا صت ہوگا اوران بیشن واجب ہوگا۔ 

کل اخترف چ مو ےکر وجب ضان کے جوانے سے او راچا مکار کے اعتبار سے وگ رم کی کے یک تر ے 
اس لیے رن می بھی اس اختلا فکو جار یکردیاگیاے۔ 
واا ری اب ين تيه او ین ان له صَیْر او عبد له تاجو ن علیہ از ئ الاب إوفرر شَفقیٍ انل 
طرفي الْكَقْد . 
رچه: اور جب باپ نے اپنے پاک رن کو لیا یا ا سے چو سے چے کے پا رک لیا ا اپنے ایی ٥ا‏ خلام کے پا کی رکولیا کی 
7 ضرت مولو جات ہے کین کمال شفقت 1 وجہے با پاد وآرمیوں کے در ے میں اما رلا ہا ےگا اور اس عقر شس پا پک ع رت رو 
عبارتقوں کے قائم متام ہوگی جی مخ ر کے ما لکا سے ہی پا تح روخ تک نے میس مو ےلپ ابا پ قد کے دوفوں طرفخو لک والی ہوگا۔ 

فوفورہ جو )ق شفقت € رارم وی پچ ذ دا بنا۔ إطرفی العقد معا ےک دولوں جاب۔ 

ہی رکا رم دول رک ے: 

صورت متلہ یہ ےک ہاگ رص رکے ما لوقو و ا یکا باپ اسےۓ تی پاک رئن درک نے با اپنے دوس رےم رٹ کے پاک دک 


7 ادا جلر(م) AREER DSTO‏ رشن اد کروی کےا ام دنا چا 
سی ی سیت ہوٹے ان یل سے برصورت می جن جا ا ہے کیونک تر کے مال اور 
ا لی چان پر با پکیشفقت سب ے زی دہ موی ےن ار ورو ی رتشن اض کا 
ایاپ وول دوفو اوا ماج ےا کے اگ رصن ر کے ما لکوازخود پاپ بی فروخ تک کے خر پر ےا درست اور ہا سے 
اور با پکوختقد کے ابجیاب وقول دوفو ں کا والی قر ار دیا جا گا اہیے کی رہن ںی با پکواریجاب وقیول دونو ںکا وای تر ارد گر 
رخ کو درست اور چا تق راردیا جا گا۔ 

رز زتهت اَی من ديم ار ِن هين از رڪ عي لا بن اينم يڪي ليم علي لم تخر لانة رکیل 
محص وَلوَاجد لَایَتولی طرفي الف في ارهن ما لَاَتَوَلَامُمَا فى الع وَهُوَ صر السَفَقَة قَ يلع 


7 ر ےد رد 


الْحَقِیْقة في حَقّه الاق له بالاب, وَالرَهُ من ابه الصغير وَعَبده التاجر الذي ليس عَليِ ڏين بمَنزلة الرَهْنِ 


من تفیهء بخلاف ابه الگبير ايه وَعَبْدِه الذي عليه دين نه یه لبهم ؛ بخخلافِ اويل باليّع 
اذا باع من هو لدي لله متهم فيه» رل تَهَمَة في الرهنء و له حح وَاحذا۔ 
تنجد : اور اگ یھی نےص یر کے ما یکو اپنے پاش دک رکھا یا ان دولوں کے پاش درکھایا م ےکی بل ےوش م کے اس 
کی نے رہن رکھا تو ہا یں ے کوک دی ویلک ے اور ایق رک میں عقر کے دونوں طر کاو ی یں ہوکنا جاک ہن 
کے دونوں طرف کا وی یں ہوسکتا اور وی ماع الشخقت بھی ے اذا اس کے ہن میں تقیقت سے عرو ل کٹ کیا جا گاء اور ا ہے 
یھو لے سے اورا سے اس تا تج غظام کے پا س رہن رکا نس پھر تہ ہوا پاک دک رسک ےکی رح سے۔ 
0 ۰ کے کے کان رم ےشن 
ہے اور برخلاف وکیل پا کے جب اس نے النلوکوں کے پات رمو نکوفروض کیا ہواس لے ےک دہج می لم ہے اور را میں 


بت 


کو تہ تنئیس ہے کیک ری نکا ایک یم ہے۔ 
اللغاث: 

لإارتھن چ رن رلھنا_ إقاصر الشفقة إو شفقت کی - لال ب تیاو کی جاۓگا۔ متم فيه بج 
ست ہو۔ 


وی کے لیے ایا رن خود رک ر 

صورت متلہ ہے س کہ پاپ کے ےت ازخووم نر کے ما یکو رہن رکھنا چا تا ہےء اک طرع ان تیھد لے سے اور اپنے غیر 
مقر وش ماج کے پا کی رن رکھنا چائز سے مان اکر کی ا اکرتا چا چائزنیں سق داو خود اچ پاک وک می رکا مال رن 
29 اور دی اہ فی راورعبدتا جم شی مرن کے ای ہکا سے نیز وای شی مکی بر دن ہواوروداس د ین کے م 
کے پا ںکوئی چ رین د کے بھی چات یں ہے ہوک ان میس سے جرصورت میس ایک یتک عقر کے دونو ں طرف ق اباب 


و ناب جریم جو نہر BRERA‏ رشن او کر دی کے امام دسا جا 
ونبو لک تول ہون لاز مآ ربا ے ج کرک وا رکا عقر کے رولو ں طر فک مر رست ن ہے اور باپ ےک مس ہم نے 
ا تقیققت سے مرف اس سے اعرا کیا س ہک با پکی شفقت دحبت ای در ےکی ہوٹی سے اود اس می ں نظ راو رعنایت والش ت کا 
پھلو الب ر ہتا ہے لہا با پکوخلاف تیا ی قد کے دونوں طر کا متولی ہنا لیا گیا سے او رآ پکومعلوم بی ےک ماثبت علی 
خلاف القیاس فغیرہ لایقاس علیہ ن ج چ ڑ غلا ف تیا یں خابت موی ہے اس پر دوسرکی ہی کو قیا کی سکیا جا جاء اس لیے بی 
واس یس با پکا درجرادرمریت یکین دیا جا ےگا اور پھر پاپ کے کن بس ہے عالت معدوم ہے اس لیے اس جوانے ےکی وی 
کے می تقیقت سے عدو یی سکیا جا ۓےگا اور چوک این ھراو رحب ج خی مقر ون بھی صو ولا ی کی وجرے انان کے اپنے 
2 کے در ہے مس ہوتے ہیں اس لی صورت میں جوم و کیا ے دای اس کک نر بے اور خلا مکا بھی سے۔ 

بخلاف ابنه الکبیر الخ ایک ممل یسک اکر ی سن رک مال اپ با ود بے کے کے پا رین دکتا ہے یا 
اپنے تارف شروش فلام کے پاک رکا ساو ہہ درست اور جا سے ؛کیونکہان دونوں و یکوولا یت مال یس سے لبر اہے کی کی 
رح مو گے اوراشڑچی کے پاک رہن رکنا ہا کد ہے اس لے ان کے پا بھی رہن رکا ہا کد ہوگا کن کے ان ےکی جاترس ہویء 
چنا تچ اکر کی ان لوکوں میس ےکی کے ھرس رکا مال فروخ تکرتا ےا ہا نیس سے کیونکہ ای کک می ہمت سے اور بھی سے 
دام می فروخ ت کر ن کا الرام ہے الہقہ ان کے پاس رن کے کوٹ تہس ت یں ہے یوک رک نکیا عم ایک بھی سے اور ووی ۔ 
اسیا ہکا نموت ہےء اس لیے من رکنا ہا تد اور تکی دجہ سے کے مت ہے۔ 
ران اسْتََان اوّصِي لیم فی سوه مامه فَرََیَ به ماعا ْم جَازَء لن اة رحج 
وَالرَمَنَ یق ءا لِلْعَق قيجوْز» وگذلك لو ِتَجر لم َارتهَنَ او رَھَنَء ن الدولۍ لَه ايجار تغمیْرا 
لمال اليم قَلابَجدٌ ب من الارتهان رالرهنء ل ایفاء ء واستیفاء. 
رچه: اوراگر کی i‏ کے کے اورا کےکھانے کے یفخ ل اور اس کے ےس شی کا وی سا مان رک ن رکھا ‏ چان 
ہ کیل ضرورت کے تت قرش لین ہا کے اد رکآ دی کے لیے ہوتا ہے ای لیے چا ہےہ ای طرں اکر کی ےم کے 
تا تکی اور رک کان دی کیا( تو بھی چا تد ہے )بوتکم کے ما لکو بصا ےکی خوش سے بھی کے لی تیارس یکر انل 
ہےابرادو ران لے اوردینے سے پچھلکا راا پا ےکا یوت یرد ینا اور لیا کت 
اللغأث: 

مان 4ش لیا کسر ة لہا شاک اجر پا تار تکرا- - مر ر مال بڑھانا ا 

ٹیم کے رض کے بد لے رین ن ارکھتا: ۱ 

صورت لہ یہ ہ ےک اریم سی کےکپٹرےاورکھانے کے لے کی ہر ترش نے نے اور اس قرش کے وش دوج موی 
امان دنن مرکو د ےلو ہے درست اور جات سے کوت ھا او رکا اما ی رورت کل ے ے اورضرورت کے حت قرش لین چا 


1 نال جلر 9 EEA DAES‏ ران او روک کے احا وما ی ) 
ہے اور وہ رن کےذر ہے ا رض کی وای موی ای لیے دی کے لیے شی مکا سا مان رن رکھنا بھی چا تا ےکوی کی خرن 
کے مطا لے اورت ی سے فوا ر ہے اور یکی ۔ 

وکذلك الخ اکا مال ہے ےک اگ ہی سیکا مال بڑھان ےکی نیت سے تھا تکرتا ےا ہے ایی بات سے اورک یکو 
ای اکرنا چا اور ار دوران ارت رن لن سے الوت ہا ےو اس ےکر نی ںکرنا جا ےکیون پار ت اور سان و 
یس رن رک اور لی ےکا معاملہناگمز ہے ہے اس لیے کی جا سے۔ : 


وو رہ ےہ وو در دو کو ع۶یں ‏ رل 


رس ےج ررر شاو ےے۔ْ۔ 3 سک ےم : 
وإذا رَهَنَ الاب مَتاع الصغیرِ فادرك الابن وَمَاتٌ الاب لیس إِلابنِ ان یَرده حى 
اا ان اذ یف الب ریت ل قاع رف مه ازل غ لوا ا 
لازما من جائبہء اذ تصرف الاب بمنزلَة تصرفه بنفيه بعد البلو غ لقيامه مَقامَة . 


j) 


3 
ا 
” 


ےآ در و 
يقضي الذين لوقوعه 


ترتجد: اور جب پاپ نے سی یا سابال رک رکھا ہو اورصخر ہام وکیا ہواور باپ ھرگیا نے کد یق کین س ےک وہ مہو نک 
ول لے بیہا یک کک د ین ادا کرد سے ینہ ا لکی طرف سے دان لازم ہوک وات ہوا ہے ای ل کہ با پک تصرف چ کے 
ال ہونے کے بح رودا کے تصرف کے در ہے شل ہے یوک باپ چک قائم تام ہے۔ 
صن رکا رم نکی ےھ ےک ؟ 

مور سل ہے س ےک اگ ری کر کے پاپ نے ص نر کے دبین کے جون سس راکو سا مان رہن درکھا تھا اور ہاگ ہونے کے 
بعدوول ڑکا اس ساما کمن سے ینا چاہتا ےن عم ہہ ےکہ پیل دوھک کا دن ادا کر ے٢‏ اس کے بعد اپنا سا مان نے »خا پاپ 
زندہ ہو یا گیا ہو ہکوہ بلوغت کے بحد با پکا تصرف ےکا اپنا تصرف شا رکیا جات ےگا اور تصرف لازم موکر وا ہوا ےء ای 
یے مر کان د سے سے ممل میس موک ۔ 

وائ دس ےک عبات میں و مات الأب کی قیرقیر انفاقی ہے او راگ باپ زندہ موت بھی ب آم ے۔ ( ای تل ) 


ری 2 اھ ہےے وج دوہےہے و 2 کک ود 3 لا 1 2 
ولو كان الاب رهه لنفسه فقضاہ الابن رجع به في مال الابء لانه مضطر فيه لِحَاجَیه إلى إحيَاءِ ملكه 


ح۲ 


سس 9۶ ود ہےے۔ 


فاشبه معیر الرهُنء ودا ادا َلك قبل ان فتك ن الأب بَصِیْر قاضيا ديه ماله قله ان بجع عَليه . 
زچه: اور اکر پاپ رک ال فود اپ رش یل رہن رکھا مو اور ہے نے ا سکا رض ادا کروی ا وہ اسے پاپ کے مال 
سے دابل سک ؛کیونک کا اپٹی ملک کے احیا مکی تقاط راسے ادا مکرنے پ مجبور ہے ہلیذر اہ ممیر رک کے مشاہ وکیا اور ا ہے تی اکر 
بے کے ا کو ترا نے سے پم م ہولن بلاک ہو جائۓ ای لی کہ باپ٭ ہے کے مال سے اپنا ترادا کر نے دالا مرگ ار اٹ 
کو پاپ نے وایں لک ےکا ہوگا۔ 
اللغاث: 

ضر 4 بور إمعیر الرھن ر نکوعار یت د ۓ دالا۔ فلابیفتکہ پ4 ا سے بے _ 


3 نْا با جلررم) 6 1 کر ERA‏ 5 رین او کروی کے ایا وس کل جا 
اکر ما پس رکا مال ان قر کے بے ر ر کے: 

صر ست یہ ےک اکر کے باپ یکا قرضہہواوردد با پم خر کے ما لکواپنے تر ےک کک رکددے پچ بدا 
مک دول ڑکا اپ با پکا تر ضر اوا یکر کے اپنا مال را ستو اسے بین ٢وا‏ کہ دہ اپنے باپ سے انتا مال ویش نے نے جت اواکی 
دن ٹیش صرف موا سے کہہے ما لکووائیل ےکر اس کے ذ ر ب تچارت دخ رر نے ےکاحا نع ہے ادد ےکا م دین اا 
کے بی اکن ہے انس اک ادات دن کے لییے الا با پک اجازت ہوک ن دلا ا کی طرف سے اجازت موجودے 
ای لیے ےکا سے باپ سے دی نکی مقار بق ر مال وای لک کان ہے۔ 

اور بر سبل یر رن کے مخابہ سے ز بی ےکر ےق رض با جیا نج کے پلک اس وقت رو ےکس تھے اس کے 
اپناکوکی سامان زیر دی ادد کہا کہ یسا مان رن رکوکرقم الد سے دوہی رادار لےلو چنا نچ زی نے خالد سے دد ہے ےل چ رر 
نے مال دکا د ہن ادا کر کے وہ سامانع لے لیا تو ا بج رکو بین ہ ےکر وہ زیر سے دین کے بقزہ روپیے وصو کر ے ا یکوفقباءکی 
اصطلاح یل مج ر رک ی رن عاد یت پد سی دال کہا جا جا ہے :فو جن سط رح مر رین مد اون سے وایکں یکا کن دار ہے امے 
تی صورت ملہج بٹابھی باپ سے رق لین ےکا ن ے۔ 

وکذا إذا هلك الخ ا یکا ماگل ہے ےکر با تق ہوگیا مجن اھ اس نے مجن سے مہو کو رواب نیس تیک 
رمو ٹن کے قیضے ٹیس جلاک ہ گیا تاس سورت میں کی ہیلک اپنے باپ کے مال سے قرف لک مق رار مال وصو لک ےک یوگ 
ال صورت میں کی ہلا کی مرہون سے با پک تقر ضاداء وکیا لپا س ےکوال سے وائیں ہکات ہوگا۔ 
ول رَه دين على نا تقر یکین على اکور جا رلاشیتاله على اَی زی وان و 


6 ا 


سر تی وت سو ات أب الب اذا 
کی اٹ أو رصي الٗب. 

تنجد: اور اہ پاپ نے اپنے اوری٥‏ خی پلا زم قرش کے کون رک مال رک رکعا و ہا ت ےرگ بیدوجائز چچززوں پتل سے 
چم راک مرون ہلاگ ٢و‏ جا ےو پاپ اس یش سے اہپینے صے کے ابقدرلڑ کے کے لیے ضا موک ؛کیوکہ اس نے ای مق دار یس اس 
کے مال سے اپفاد بین ادا ءکیا ے اور ا ےی دی ے اوا ےک داداہے ج بک باپ ابا پکا وی ٹہ ہو- 


ا او رر رروں کے مو کشر کے می دنن : 
صورت ستل یہ ےک ار کی صفیر کے باپ پر دوسر ےکا ترش ہواورخودائ “یر کی اس دوسر ےکا ٹرش ہواور دونوں 


رضوں ےگ با پخ رکا مال رین رکد ےا یردرست اود چائز ے > کیرک ہے دوجا اھر تل ہے اور اگ رصرف باپ پددین 
ہوا با صرف جر پردین موتا اوراس ایک دین کے وس با پخ رکا اماك رمع دنا تو پار ہوتاءلبذراجب اس نے دوقرضموں کے 
عیٹس ا سکا بال رن کی و کی چان ہوگاء اور اگ رم ہوا موجن کے پا کی ہلاگ مو ہے نو باپ اس حص دین کے بت رسن ر کے مال 


0 نا بای DBT ESRD!‏ ور جیپ بک رین او کی کاخ کک جا 
کا ضا کن ہوگا کیوئ ہس رکا مال باپ اورک ر دوواں کے تر تے کے کو رک رکا گیا ے: ای ےکر کے مال سے اس کے دی 
کے رتو ساقط ہو ہا ےگا ابت باپ پر کے لے اپنے حصہ دین کے بز ران واجب جوک ای سل ےکہ باپ نے ای مقدار 
میس شر کے مال سے ایفاد بین ادا کیا ے۔ 

وكذلك الخ فرباتے ہی ںکرصورت مت شس جوم با پکا ہے وی ٹیر کے دادا اود وی کا بھی ہے نی ننس طرخ پاپ 
اپنے دین کے بتر ررر کے ما کا ضا کن ہوگاء ای طرع ہنی اور دادا کی ضا ی موں گے_ 


ای 3 


رز رن الي تاعا لم في دين سم عليه وقبط ارهن ثم ره لص اج الم قاع 
في بد الي قا حرج من الرَهُن وَقَلَكَ يِن َال الي ن فل لصي عله يتفه عة اوغ 9 
ِستکَارَۂ لحا جة الضَّيٴْء الحم فل هذا على کا نة رن مَاء الله الى 
ترڑچه: اور اکر ھی نے یم کےساما نکی ایی ے قرش میں رن رکھا جو ای نے م کے ےل تھا اومن نے مرہون م مہ 
کر ری نے گی مکی ضرورت سے اس ھرہو نکو من سے تیار نے لا اور وہ کی کے ہیں ضا موی ووو را سے 
مار وکرم کے مال سے بلاک وکا ای نیک وی کال بوفت کے بعرم کٹ لکی ط ر ہے کیک بھی نے مرہو کے 
کی ضرورت کے نی مستعارلیاتھاءاوراس میں بیجم ہے ا تعمل کے مطا بی سے چم ان شا ء اللہ ہیا نک یں گے۔ 
الات : 
طاستدازہپ فرش اگنا۔ استعار 4 عار یت طل بکرنا۔ خلاضاع 4 ضا ہوگیا۔ 

اکر یکا رکھا موا رن جلاک ہو جاے: 

مورت کہ ریہ س ےک کیا ےکا با پنیس تااورمرنے سے عل ا کی حضاشت باپ ےکی بھی کے سپ ردک تھی یی نے 
ےکی رورت خلا طعا م اورکسوہ وره کے لے دی سے برد رض لے ورای کیو بھی نے یم کو سان قرش 
خواہ کے پا کی کن رکعد یا اود مرک ئے ای پر تنک کرای ر ہے دنوں کے بعرم وای اما نکی ضردرت درکار ہو اور بی نے 
مرن کے پاش سے دہ ابا لےلیا اددانفاقی سے دہ امان بھی کے پا ی پلاک م وکیا و اس سورت می عم ےک مک ال 
خا کیا جا گا اور ای کی ہل اکر تیم کے با کی پل اکت ہوگی کہ مالی ھرہو نکی اور مر کا قر ضہ ہرستور پات اود برق رار ر ےگا 
کیک وی نے ےکی ضردرت کے لیے متا مرہو وتوا ر ہا تھا ادر چوک وی کل م ےن یس ایا ےجیک بلوخت 
کے بعرم کا انال ء اود اہر س کاک رخ وویم اغ کر اپنا سام نی کے پاس رن رکٹ پرا کی رر ہے اس نے لتا 
یتو ا لت لا و ات تی رت نز من موہ پل لکت یم کے مال 
سے کی شارکی جات ۓگی ارما کا قرضہ بدستور با ر ےگا -( کا ) 


3 


و - یا ر( رو س ےھ 2 2 
وَالعَال دين عَلّى الْوَىِي عَعَْءُ هُو الْمَطَالّبٔ به ثم َرْجِم بالك عَلّى عَلّى الصّبيء »لاه عير معد في هذه 


22 


7 نایا جلر(٣)‏ ۹ 1 TABLA ED‏ 07 و ي 


¢ 9 ا 


الاسَتعَارَة ِذ هی لاج الطٌِيٰ: a‏ لله مته اذ لَیْسَ له 


الاستَعُمَال في حَاجّة نفِة. 


تنجچہ : اور مال وی کے او ررش موک ا سکا مطلب بی ےک وی بی سے اس رخ کا مطالہ کیا جات ےگا و رفاو ۱ 
ے سے رجو کر ےگا یوک اس استعارہ بش دہ رکیل ہے+ اس کہ مہ استھارہ ست ےکی ضردرت کے لیے ہے او راگ کی 
نے اپنی رورت کے لے مستتعارلیا تھا نو وہ چے کے لیے ال ما لکا ضا کن ہوگا ہکوہ دہ رن ہے اس س ہک ای ضرورت یل 
اتا لر ےکی ولایت یں ے۔ 
للات: 
ظا مطالب بہ کا مطال ب ہکا گیا ہو۔ ڈآغیر متعل ا تھاوز نکر ے والا۔ فڑالاستعار ة عار یت بر لتا 
یروضاحت: 
ستل ال سے م بوط ہے جن کا ماگل ہہ کور تیگذشہ می جب مر نکا دن بائی ہے آ خر من اوردائ نمس 

سے اپٹاد ہن وصو لک ےکوی سے یا م ے؟ ای کے تلق فرماۓ ہی ںکردائن وی سے ا دی کا مھا کر ےء کیوککہ یھی 

نے تی اس سے دی کی لیا تھا اوراسی نے بی ھرہو نکو وا بھی لیا تھا اب اگر یی نے دہ دین اور چرم ہو کا استعار و تیم کے 
لیےلیا تھا تو وہ دی نکی مقددار ما لکوم سے واب نل ےگا یقت N‏ ےکا پر مان واج بکیا 
جاۓ اوراکر ای نے اتی ضرورت کے لیے درن یا استھار ول تیان جرد ر نکی مق دار ما لکا وہ م کے لیے ضا کی موک یوک اب وہ 
تع ری اور رش ہے اورم کے ما لیکو بی ضرورت میں استھا کر نے والا ہے مال اک اسے ا یکا یں ہے۔ 


ولو عصبه ص اض بد مار هَن فَاسْتمْمَلَ لحَاجَة تسه تی فَلَكَ عند لوي ضَایِن يمه لاه معد 
في حَقِ المرتَهن بالْعّصب وَالاسُِعمَالء وفي حَقٌ الصبى بِالْاسِعمَال في حَاجَة تفه فَیْقَطی به ادن إن 
ہے5 ہے سو ر 


گان قد خَل فان کانت قَيمَتة مل الین 8 الى الْمرَتھن وَلَاَرُجع عَلَی لبم 30 ج للم لی 
020ھ جب له على اليم فاقيا قصَاصًّاء وَاِنْ كانت قَيمعَة قل مِنَ الذَيْن ای قَذر الْقِيمَة الى المرتَهنِ 
ادى الإيَادَةمِنْ مال اليم لئ الْمَضَمُوْنَ عَليه قَذرالِْيْمَةِ لاعَيْرّء وَاِنْ كانت قيمة الرّهُن اکٹ مِنَ الین 
دی قَذر اَن إلى ارهن وَالكضل لِم 

شید ور کر زین کے کے مو ن ھی نے فص بک نے ایت مین سکیل رن ا ان جک مرن وی 
کے پا بلاک ہڈا می ا کی تب کا ضا کن وکا کیک وو مرون کت مس قصب او رانا لکی وج سے ری ہے اور کے 


POLES AERA ہر‎ Sr ai 
کے میس اتی ضرورت میں اتا لر نے 01 وچ ہے تحدکی ےلپ ذا ال کے ڈ ر چ د ین ادا کیا چا ےگا ارا یکی ادا کک وفك‎ 
آکیا ہوگاء ناخ راگ رم ہو نکی ھت دن کے برا ہو ای اسے مرک نکودید ےگا اورشیم سے پچ بھی والہ یں ےک کوک یم‎ 
کے وی اتا ی داجب ہے متا کی کے لے یم رواجب ےل دولوں ٹیل پام منقاصہ ہو جات ےگا۔‎ 
وان قبت درن سم ہو یی آم تکی مق داروم ہین کے خا ےکردے اور چو بڑ ے ا ےم کے مال سے اداء‎ 
ا کی برع ہو نکی تمت کے بترن یشون ہے ت ہکہای سے زیادہ۔‎ 
اوراگر رک نکی تمت دی سےزیادہ مولو وی رین کے یرم نکوادا مک ے اور جوزیادہ وو ب‎ 
طڑالغصب ص بکرناءن ہا تر دائ ۔ حل قر کی ادا یکا وق تآ جانا۔ و التقیا قصاصا 14 یں میس برای رای‎ 
۱ ہگ‎ 
مرکوروصورت میں وی نے اکر را یوفص بکیا ہوڑو ایک م:‎ 
صورت ستل یہ ےک ھی نے من مکی ضر درت کے ل ےکی ےق رض لیا وای کے پا جم کا سا مان رن رد یا ء اس کے‎ 
بعد وی نے ال ساما نکومرن کے پا ی سے فص بک رلیا اور اسے اتی ضرورت میس استعا ل کر نے لگا ہا ںک یک دوسا مان بھی‎ 
کے پاک بلاک کیا تو وی بے اس ساما نکی تم تک ان واجب ہوک وکر ای نے مرن اورم دونوں ےت میں ز یادکی کی سے‎ 
مرن ےت میں ذیادف ت اس رح س کاک نے اس کے پاش سے متا رمو نکوخص بک کے ا ے استعا لکرلیا اور ی کے‎ 
تت یں ذیادثی اس طود پہ ےکی نے اس کے ساما کا ی ضرورت میں استعا کیا حا لاہ اسے بی یں ہےہ ان زیادتوں‎ 
کے ازال کے لیے وی بر متام رمو نکی تمت واجب موی اور اکر دن کی ادا وت آ چا وک و ای سے مرک کا دن ادا مکی‎ 
جا ےکا سکیل تین سور ہیں:‎ 
پ8 اگردین شلا پان و(۵۰۰) ک ہواورمرمو نکی تمت کی پا سو(۵۰۰) سی ہو یی وہ تمت ھا کے مر نکورے دے اور‎ 
معام لصاف اورکیت ہو جا ۓگا اور یکو شیہم سے کی چ کا مطال ہکات نیس ہوگا کیرک اہ چہ بظا ہراس نے سیکا دن اداء‎ 
کیا ےکر اسے اس نے ابی ضرورت می استھا لکرلا ہے اس لیے جم پہ ٹا ہی کان ہے اسنا عی استعا لکی دجہرے بی‎ 
کے ق نکوادا مک ردیا ہے اس یے اس ےک میں شی ماد و نبھی اداء وکیا چراستمال‎ i ا ے اور چوک می‎ 
گی دجرے کی پر داجب ہوا تھا اپا وولوں طرف سے حاب صاف اور پرابر ہے اورک کوگھ کی سے کے ما گے او رمطالہہ‎ 
کر ےکا عق نکی ے۔‎ 
)ہو‎ ٥۰ ( دوس ری رت ہہ س ےک ہاگ رم ہو نکی تمت دین کم ہو لا درن پاچ سو(۰۰ھ۵) جواورم مو نکی تمت چا‎ 
)انی حب سے اوا ءکمر ے جود کی تمت ہے اورس(٭٭۱) رو ےم کے ال سے ادامر ے ہو‎ ۳*٥ ووی پارسو(‎ 
بھی نے مرمون کے تلق زیاونی کی ےلپ زاای مر ہو نکی ہی تت واجب ہوگی خوام وہ ون ےم مو یا زیادہ-‎ 


7 003 جلر(م) EDED‏ ا ا ران او کروی کے اکا دس اتل 

چ تہ ری شل ہے ےکم ہو نکی تمت دین سے زیادہ ہو ا بم می کرد ین کے براب رت کی مرن نیکواداءکرے اور جوقزیادہ 
ہواسے چپ چاپ دای ہا تھ ےش کے جوا کرد سےا کہ جن ہک یکی صورت می ہی کے مال سے ادا ھی ہوئی 
ےا ٹاہ ر ےکہز یادلی اصورت یل ہز یوی یم ی کےکھاتے میں جات ےگیا۔ 


0 و وروہے_ بسا وو ےوک ڈرں کی ب 
تی الین وة رهن شش نی سر حو الحرم س جنه ف 


3 سب سپ 3س و 


حل اَل كان الْجَوَابُ عَلى التفُصیْل الذي فَصَلنَاه. 

تنجد: اور اگ ادا دی یکا وت نآ یا ہو مت رن موی کرت کی مجن کے و کر موو کر ےکی وجدےاکیا 2 
لضان لاا ی کے پاس تمت رہن موک یھر جب اوا یکا وت تآ ےگا ت ہا ری بیا نکردہفصیل کے مطاب یحم ہوگا۔ 
تل کک وشاحت: ۱ 

ا کا عا لی ہے ےک کی یس ادائین درن کے حا سے میا نکر دہ ہمارکی ت م فیلات ای صورت رگول ہیں جب 
ادا دی کا وق تآ چک ہو کین اگ رابھی اوا کی دم ن کا وت نہآیا ہواوراس میس رتا ر موتو ا صورت میں مرہو نکی قبت مرن 
کے پاک پھر سے ران ری جات گی کیو قعص بک کے ای نے موجن ک ےج نتر مکوفو کیا ے اور تست چوک مہو ن کا برل 
ہے اس لیے مہو نکی ط رح اس ےبھی مرن بی کے پاس رکھا جات ےگا اور جب ادا دی کا ون تآ ت ۓگ نذ انل میس پیا نکردہ 
تتعبلات کے م طاق ادا یکی جات ےکی _ 
راواه عضب وَاستَعَمَلَه لَحَاجَة َة افير حتى ھَلَكَ فی دہ يمه ق ارهن وَلا َلايَضم ت۰ت 
۹ اسشا اجه الشیٹر لی بکزہ ركذ الف َ4 ولاية أذ مال اليم ؛ رَلهٰذًا قال في 


5 وع ت کے سے عو دی 


الافرا ر اذ ا 


۲ 


تي 


اخ اا لَك فی دہ 32 َضَمَتة للمرتهن ياخذۀ بدییه ِن گان قد حل يرجم ِي عَلی الصَعبْر ن 
لیس ب نخد بم تل ُو ال وان گن تول کون رم عن سس رت ٹہ 


ہے5 


وَيَرجع الوَصی عَلی الصبي بلك لما رتا ۱ 

تنا : اورک یی نے مرہو نوفص بک کے ا ےک نی رکی ضرورت میس استحا لکیا یہا ںک یک مرہون ھی کے تی می لاک 
ہوکیا تو ی ہن مرن کے لیے ا س کا ضاصن ہوگا کین ہن غر کے لی ضا نیس ہوگاء اس لی ےک یح رک ضرورت میں مررمو نک 
استعال تدر یکیس سے نیز لین بھی تعدیننیس ہے »یوک وک یکو شی مکا مال لی کی ولا یت عاصل ہے٠‏ اک لیے امام حھ ول نے سوط 
ک تاب الاق را بی فر مایا ےک اہ باپ ا کی سن رکا ہا ل غص بکر ن ےکا اف را رک یں تو ان ہے نیس لا زم مرکا کوک (ا نکی طرف 
سے ) فصب متصو ربیل ہے اک سل ہکان شی سے برای کے یسر کے الکو لی کی ولا یت عاصل ے۔ 


0 آ الہاے جلرزم) SERAD ٤‏ ® و رشن اورگروئی کے انام وسا ی بر 

بر جب رون بھی کے ت ٹیل بلاک ہوجاۓ لو دی مرن کے لیے ایک ضائکن ہوگا سے مرن اس دن ےنس 
لگا امہ دی نکی اوا جن ی کا وقت مکی جوک اور ھی غر سے اسے وای نل ےگا کیرک وی تحر ی کنا ہے بلک چ کے ےکا 
کے والا ےء او راگ اوا جک یکا وقت نہآی بوت دومن کے با کی رن ہوگا یھر جب ادا نکی کا وت بوگا تو تن ای میں سے ابا 
دب نے لگا اور وی اس سلسلے میس بے سے جو کہ ےگا اس دک لکی دجہ سے سے ہم میا نکر کے ہیں۔ 
فصب کے بعد اگ رم یکی ضرور یات یس ہی استعا لکیا: 

صو رر ستل ہے س ےک ہاگ مال ھرہو لوی نے من کے اک ےغحص بک ر کے ا ےک رک ضرورت میں استعا کی اور 
وہ مال وی کی کے قتے سے بلاک ہوگیا نو یہاں دی پرصصرف مرن کے لے تان داجب ہوگا اورسنجر کے لیے طماان واج یں 
ہوگاءکیوکہ اس نے ارہ مرہو کو رکی ضرورت اور حاجت ٹیل استتعا لکر نے کے لے غص بکیا تھا اور ہے ا یکی طرف سے 
تحدکیکیں ےک مو جب مان ہواور٥‏ خر کے لے مان واجب نہ ہون کا مطلب ہے س ےک جب بھی من نکو مان د ےگا تو ال 
ا قرا رک نی رے واس ےک ج گال ے لے وای مورت میں ہی کور ے رجو کا یں دیاگیا ے وتک وا ںاور 
م کے یکی یھ یکو ضامکن بنا گیا سے ۔ 

و کذا الأخذ الخ ا کا اکل ہے ےک ورت متلہ یش دی بر صرف مھجن کے ان داجب ہوگا اورصخیر کے لیے 
تو تو وت 

4 استعا لکر ےکی وج ے وی پر ان واجب ہو_ 

لا نرکا بال فص بکر ےکی وجہ سے اک بر طمالن واجب ہو- 

یددوضصورٹیش ہیں اور یہاں بیردوفوں معدوم ہی ںکیونک “نر نے اس ما لکو اہین ذالی کام نمی استعا لکیا ے بی نی ری 
عاشت میں استعا لکیا ہے اس لیے اس ہوانے ےآ مان داجب ہو نے سے ر ہاء اور دوس کی صورت ال لیے معدوم ےک م یکی 
طرف ےن رکے ال غص بکر تق یں موتا ؛کیوک یی رکا مال بھی کے لیے ما رہتا سے اوراسے ےکا باقن دار رتا ے٠‏ 
ای ہے امام مھ ولچ ے سو کی کاب الا راد میں فر مایا ےک اکر اور مک باپ با ا کا کی اس کے ما لکوخحص بک نے کا 
اقرا رک بی نے ا کار اترک ہوگا اور ای اق ارکی دج سے پاپ جا یی ےےل زم کی ہوگاءکوکلہ جب یں ہمہ وق مخ رکا مال 
ل ات ہے کو 9 خرا نکیطرف ٤‏ وکا و چب کی ور رای جور اور 
فصب کا نا میں دیا جات ۓ گا بعال اس جو انے ےکی کی کسر کے لیے مال بعتا کا وجب ساقط ور ہا ے٠‏ او رصرف اى 
ن کے د بین کے اپقرر بال واجپ ہوگا اور انل مین با نکردہ چیا ر یتیل ت کے مطا یی دی نکی ادا گی ین یی 
ك فاذا هلك ہے ےت سن کے 


سے بر حر 3 ر ر 53 8< 


تنجد: تحت 


0 آنٴاہی © ۰مھ OER SL‏ 1 تع 
ہے لزان بل سے چ رای چ رئ کال ہوگی۔ 
درامم ودنا رکا ر“ درست ے: 

رہ کا ق دراو یر سین ریا وٹ ہےادددراہم ودنانیراد کی اوروز ف ہچ ے اسیا نف ہوم ہے ال ان 
ٹس سے ہر کور ن رکا درست اور چا ے۔ 


ان رُهنَث بجنيها گھَلگٹ َلك بها مِنَ الڈیْن إن حلفا في الْجَودةء نه مغر بالْحَوةَة عن 

المَقَابلةَ بجنسهًاء وها عند أبي خَيیقَة ياي »ن عندة بَصِيْرّ مُستوفيا باعيار الوزن دون اليم 
E‏ 3 ص 

وَعَندَھْمَايَ : َضَمَنْالْقِيْمَةمِنْ خلافِ جنه وَتکون ر مکانة. 


ت چه: ب اکر اشیاۓ کور مکواب کش ےئپ رک دکھا او رم رہوان بلاک موک و دہ اسے شی دب کے موس لاک ہو اکر چ 
گی میں دونوں تلف ہوں مکی وہ اک کے تھے متقابلہ کے وقت ع گی کاکوئی باریس ہے اور یمم امام ابوعنینہ ولچ کے 
ھال ہے کیوکمہ ان کے ھال یجن وذ کے اقتبار سے این دی نکووضصو لک والا ہوگا ہک تمت کے اطتبار سے او رخط رات 
صا ین با کے میہاں مرن مہو نکی خلا فیس کی تم ت کا ضا ہکن ہوگا اور وہ تمت مہو نکی جکر کن موی _ 
اللغات: 

لجو د مدکی ل المقابلة ایک دوسرے کے ےا سے ہونا ستو فی وضو لک ے والا۔ 


اکر اوہ چ ڑ یں ہلاک ہو جائ یں ا نکم : 

مورت ستل یہ ےک اگ درا مکو وراتم ا دنات کو دنات کی چرکیگیلی با موز ونی چیک موز ونی یز ےی رن رکھا اور 
مون پلاک موی تو وہ ا سے ل اور اپنے برابد درن ےک ہلاگ موی اکر چ جودت اورع گی کے اعتپار سے د ہیں اور رجن مس 
فرق م وکیوککہ ج گن کا ھکس کے اتج متا بل ہونا ےا ع رک یکوک انتا رکا ہہوتاء بک ہے برایر کی حیٹ الوزن تر موی ے 
اوروزان کے اعتبار سے درام وراتم ANG‏ ہو 22 کے اعظار سے بپاھوفرتی ہوا سے ریلم اونفبیل حرس امام 
الوعیفہ جیپ کے لک کے مطا بی ے۔ 

وعندھما یضمن الخ ال کے برغلاف حرات صا شن ےت کے بیہاں کن درام کے غلا فی جس ق دنا ر ے 
مرو نک تم کا ضا س ہوگا اورسو (١٭۱)‏ دج مکی چک وہ ا ۓ دنانی را نکود ےکا جوسو( ٠۰١‏ )رر مکی مت اور مالیت کے ایر 
ئ0 دنانیرکو درا ب مکی چگ رک رکھا ہا ےک ۔ 


1۱ سھ] ٤‏ د۔ 


وی لامي الور ان ر ررق ِو ون عَتريعَشرَو تس ع هر بَا قال ند معتاه ٥‏ ان تکون 


فته مغل وزنه أو أَكَرَء هدا الْجَوَابٌ في الوَجُهَين بالاتقاقء لن لاسْيْقَاءَ عِندة باغْتارِ لوزن وَعِنْتَمُمَ 


72 آْا بل جلر(زم) GSA SPER‏ کچ رین او کروی کے احا مو انل 


بغار القَيمَّة رهی مغل الین في اول ريده لَه في الثاني َصِیْر قد الین مستوفیاء فان کات 
رزچه: اورا تر ےک ام ند یکا لوٹا رین کیاکی سک وزن دک درم ہے( اوراےے )دی درم ےشن( رن 
رگھا گیا ) اور وہ ضا ع ہوگیا تد اس چ کے بد لے ضا ی ہوگا ننس کےمیش وو رہن تحضر ت مصت فر ما ے ہی ںکہ اا کا مطلب ہے 
س کل ےک تست دی درم کے برای ہو یا ای سے ذیادہ ہوہ ہے جواب دونو ں صورتڑں یں بالا تاق ہے کیک امام ام وید کے 
میہاں استیغاء وز ن کے اخنبار سے سے اور رات صا ین کے بییہاں تمت کے اختبار سے سے اور گی تصورت میس تت دن کے 
براجہ ہے اوردوسرکی صورت ٹیل اش سے زیادہ ےا مرن داہن کے تروصو ل کر نے والا ہو جات ےگا مین گر ال کی قبت د سے 
کم ہو وہ اختلاف ڈگور ے ے۔ 
اللَات: 
ابریق فضة چ پا نک یکا لوٹا۔ 

گمش ضا بط تفر ہو نے والا ایک مت ل: 

صورت ستل بی س کک کوک مک کے عون رن رسک ےکی صصورت ٹیل امام صا حب ول کے بیہاں دزن کے اتپا ر سے 
استیفا ء وکا ج بک تعظرات صا کے ییہاں تمت سے استیفا ءہہوگا ےو کہ اع حرا کا اپنااپنا ضالطہ اور قاعر کے ےہ ای 
ضا لط شرع 7 امام وش ے مائ نر یں بیملہ یا نگیا ےک اگ یٹس نے پاند یکا لوا س کا وزن دک و رکم ہو 
دیس درم کے کوٹ رن رکھا اور مجن کے تش میس وولو بلاک اور ضائح وکیا نو ہے ہلا اکت ان دک درا م کے کوش شا ری جائے 7 
جن کےگوٹس لوٹ رہن درکھا تھا صاحب بداہراا لکی ید وضاحم کر کے ٢و‏ سے فرمات ہی سک ہاگ رواٹ ےکی تت اس کے وز ن 
یش ددم کے برابر ہو یا اس سے زیادہ ہوقو امام صاحب تھے اور صا ن دوفوں فر لی کے ییہاں برابر ہونے اورزیادہ چو نے دونوں 
صودبوں میں ب یحم س ےک ہمجن ای دی نکووصو لکرنے والا ہوجاۓ گا کیرک رب قاع رہ نرکورہ امام صاحب وای کے بیہاں 
دی کی ولا لی وزن اشا اورلو کا وژن رووں صورلؤں یش دین ن دس درا بحم کے برام سے اس لیے ان کے 
بیہاں صا بکاب دوفوں صسورتوں یل برا رم ے۔ 

او رحطرات صا ن کے بیہاں ال صورت ٹس دی نکی وصولا ی مت زرے موی ہے اور ووی یہاں مو جور ے 
چنا اگ رلوٹ ےکی تمت اس کے وزن کے برای ہو ظا ہرس کم نکو ال کا پوران ٹل را ہے اس لیے اس صورت بیس توکو 
ھک نہیں ے اور اکر دوسریی صورت ہو مق لو ےکی شبت ای کے ون ے ذ(یادہ مولو اور اش بات س ےک مجن مایت 
انان کے ساتھ اپنادبین وصو کر لگا اورت یاوق امامت موی کا مرن کول نھان واج بیس ہوگا۔ 

ین اکرو ٹ ےکی تمت اس کے دزن ےکم ہو راس می امام صاحب ولیہ او رح را صاخ کا خا ف ے چنا نچ 


72 ابا BERA BYES Oe‏ ری کے امام ال چا 
امام صاحب وای کے بیہاں اس سورت می بھی مر کو اپنا درن وصو کر نے والا شا کیا جات ےگا ءکیونکہ وزان کے اتتبار سے د بن 
اورم رون میں ساوا ت مو ور ے ج بک رات صا جن کے ییہاں لن بر دراب مکی خلا فک ہے تس کا فان واجب ہو 
اور ہے بت م رمو نکی چ رن کی جا ےکی 

هما أنه َاَجْة إلی سیق پالوژن لما فيه مَِ الضرَر بالمرتَهء وَلاالی اغیتارِ الع لان بوذي إلى 


ٹیو و بعد ر52 سس س ی 2 وص 


ربا قرت إلى التضْويْن بخلاف الجنس ليتق ابض وَیُجْعَلَ مَکاته م َمل وله أَ الْجَردَة سقط 


وا ٤‏ دے لد می 1 ر EE‏ 2 7 9 947 ت 1 : ےس9 س ص 7 کسر نکاس I‏ 
العبرة في الاموال الربوية عند المقابلة بجديهاء واستیفاء الجید بالردي جائزء كما إذا تجوز با وقد 
د دے و۶ ت ۶ج سے 


ا ا 9ہ وو 7 ر وو 7 ٦‏ 33 
حَصَل الإسيقاءُ جما ع ولا يُحتَاج إلى ُه وَلايمُكن تقضة اباب الضمَانء رنه 


نپ وکو 7 و سر بنا ھ2 تو 


2 ر 2 $ بر ے5 ت 
مُطالب ومُطالب وَگذا الإنسَان يضمن ملك نفسهء وبتعڈر التضمین يَتَڈر النقض . 


زچه: رات صان پت کی رمل ہے س ےکاستیفاء پالوز نک یکول صو رت کل ے ؛کیوککہ اس میں ھی نکا سرو ےار 
ہی تھ کا اتتا کر ےک یکوک صورت ہے ای ل ےک مفشمی الی اربوا ےل ہم نے خلا یں کے ات وجوب متا نکی طرف 
رجو کیا ا ال E‏ کی جک رگاجا کے بغرا ٦نا‏ یکا کک ہۓ۔ 

ححقرت امام ام ای کی وکل ہے س ےکک کے سات ما بلہ کے وقت اموالی ر بو ہے یں ع ری کا اختبارساقط ہوچاتا ے اور 
ری کے ینس جب رکا وو لکنا ہا ہے جلیما کہ اس مورت میس چا سے جب اس کے سات جم پٹ کی مو اور استیفاء بالا تما ا 
مال ہو چکا ہے ای لیے الکو ڑن ےکی ضرورت می کی سے الات طما نکو واج بکر کے ا ے فو نامک ن یں ےکر نان 
کے لیے مطالب اور طالب ضرورت پل ہے اورایے ہی انان ای مل کا ضا نہیں ہو اورننصبین حو ز ر ہو ےکی وچہے 
اسنا لواو ڑ تامحز رہوگیا_ 
اللغاث: 

مإ ضرر نتان ۔ مالربا) سود حیاع۔ طڑالتضمین € ضا بنا (إیتقض پچ رام ہونا۔ جیا پچ رہہ 

بڑھیا۔ الرّدي کي 
اشاف میں پر لان سے دلاگ: 

اس عبارت یی ولال سے بح ٹک یگئی ے اورصاحپ بدا صرب عادت پیل امام صا حب وٹ کےمخا لف قول ںی حط رات 
صانین ٹ ےتا کی وکل جیا نکر ہے ہیں جن سکا حاصل ہے ےک اٹل میس بیا نکردوصورت ستل یل اکر رہن لج او ےکی تمت 
دن ےمم موتو ا یکی وصولیال یکا واعد راس سی سے خلا فک سے مان واج بپکیا اء کوک یہاں د9 استیفاء پالوژ کا 
امکان ہے اور ری اسیا ء شی یکا اسیا ء بالوزن تذ اس ےکن نیس ےک ای مس مرن جور خاو ہے ا یک ضر ے بای 
ی کرای سے فرص و دس درام دپے ہیں اور وضصولیالی وآ کے درا ہ مک یکر ے ای لی ہکرلو ےکی تت دن سکم ہی فض کی 


I EE EE 
کی سے اوراستیفاء شیع کی یہا کک ے اس س ےک رعسو رر می ال ال ہوا موی پا یں طو دک ہم تن نے وس درام ری‎ 
د ےک آم دراہ مکی مالبت اور دن ورا وز ا یکا لوٹا لیا اود بچھرلوٹ ےکی تمت میں جو دو دب مم 7وت تھے ا ےکی رای سے‎ 
وو کیا پیہاں د باک لود بے ےکم من دس د رکم کی پارو درم وصو لکرر پا ہے او رم یتو ریا ہے ا لیے میہاں رورت‎ 
بھ یمک ن نیس ہے اجب یہاں دونوں صورتی تاکن ہیں تو یورم وکرم نے تیس ری اکان راو اخقیا کی اور وہ ے خلا یکاش می‎ 
دیناد ونر کو دی درک مکی تمت کے بت زر کل مان واج بک ناء کہ الس پر ران وکر نے اور اے لو ٹ ےکی چگ مجن کے‎ 
پاش رن رک دے پچ رمک کا د بین ادا ہک کے اس تست کا ما نک ہوجاۓ اور معن خلا ٹس کی کی صورت میس خایت ہو ے‎ 
ہیں ودنہ اتھاوئٹ کی سورت ٹیل نے بی اال ر ےکک مرن نے ابنا ن وضصول :یکر لیا ہے اس لیے جلاو ا یجاب مان غر ہک‎ 
را ہدکیوں اضار جا ء بک وچ ےک کرات صا نین بیو ھل نرک نموت جن کیا اورا نکو خلا ف یی ے واجب‎ 
) کیا ہے۔(کفا یشرع ۶ل پرا‎ 

وله الخ حضرت امام عالی ممقا مکی دمل ہے س ےک اموا دوہ ٹس ج ب گن کا کن کے ساتھ مقاب ہوتا ےا جودت اور 
عدگی کا اتتیار ساط ہو جانا سے او راگ ر ای گنس عر م ہواوردوسری میں ارش ہو بھی تح بل شن ہو جا سے اورصصورت مستلہ یل 
چکہ دین درا ہم ہیں اورلوٹا بھی ا یک یجس سے ہےاس لیے جودت او رح ےکی کا اتپا ر ساط ہوگا اور لٹا اکر جن حیث القیمت دن 
س ےکم ےک من حجیث الوز نت دن کے بابر سے اوراو کی پل اکت سے مجن دی نکو صو لک نے والا شا رکیا جا ےکا فرق 
صرف اتا موکد ین جیدتھا اود ای کے ۶وش عون نے رڈ ی مال وصو لکیا ےگر اس سے استیفاء ک ےشقن اور ای کے دقو کو 
ایی ہوگا کیو ہم پیل کی بتا کے می ںک اموا لی ر بو ہیس متقا بل کے وت جود تکا اتپا راڈ ہو جا تا ے۔ 

اور ایا ہے تھے اگ کی نے برل صرف ی کی لم می مہ وراتم س ےنم پٹ یکر کے ا کی جک رڈ کی درا ہم ق ا۶ے 
ای ط رب صو رر ستل بی ھی اکر جی دکی ہک رڈ ی لیاگیا ہو درست اور چان ہے اود جب یہ جا ا ہے ٠ے‏ طا ہر کنا ن 
کووصو لکر نے والاچھی ہ وکیا ہے امام صاحب ٹیڈ کے بیہا ںبھی او رخف رات صا کین کے بیہا بھی کی وہ اکر وہ استیقا کر نے والا 
نہ ہوت نو ای کت کی ضرورت ی ٹن ہآ مالک صاع قش استیفا ہک ضردرت ظا رکی سے جوا ام رکی بین ول سے 
کہ استطاء ہو چا ے اور جب استیفاء ہو چیا ےو اکا ق نیس ہوسکنا کیو ینف وجوب ھان کے ل کیا جات ےگا اور وجب 
تان کے لیے ایک مطااب (عطل بکمرنے وال ) اود ایک طالب (جشس ےطل بکیاجاۓ ) اہو نا رو ری سے اور ییا ںکوئ ی کی 
مطال ب نیش ہوسا نہ را من اور نہ ھی مین ء رہن نے ال لیے مطال ب نیش م وکا س ےک اس کے رون سی رڈ ک لو نے کو اس 
کادین اداء ہو کا سے اب اکر وہ طالب ب نکرنش استیفا کر ےگا تو اس یس ال کا ضر ے اورکون ای مانے میں بے قوف سے 
کہ اسیک او ررد لا ز مکر سے او رم نبھی مطا ل بیس ہوسا یوک رمو کے اس کے قضے میں جلاک ہو ےکی وجہ سے جم نے 
ا سے طالب ر ار دیا ے اورعطا اب مدگی علیہ کے در جج می ہوتا ےہ اب اکر م ا سے مطا لب قر ار دم نے ایک نآو یکا مطااب 
اور طالب بالغاظ دنر مدکی علیہاور دی نال ز مآ ےگا جو درس ت کیل ہے ء انل لیے ورت سل یش تن استیفا ناف وت ہے 
:دنق مان پلا فیک سے شا کاو جوب درست ے کیوکہ جب ہم نے ہل اکت مرو نکی مناء بر استیفا تق مان میا ےآ 


7 ناب رم DSTO‏ جیب اک رشن اد کر دی کے ا ام و سال چا 
گیا م ران یکواسں مرمو نکا ا لگ مان لیا سے اب اکرش اترا وک ر کے ہم مرن پروان واج بک تے میں کو کمن پا کیا 
ای لیت کے لیے عفان واج بک ے ہیں ھالائنکیہانسان ای ی ملک کے لیے مان واج بکرن حال ہے اور جب مان واج بکرنا 
مال ےتوب استینا کون ڑ نا کی یال ے ای لی صاحب پرایے نے انرم بکپارت دد کی ے وبتعذر العضمین یتعذر النقض۔_ 
ر وھ ہے کر گر ض ووي وس و ا کن رض کا وا وی ما سے و فو وو د 27 ث 
َيل دم عة مادا اسْتَوقَی الزّرْفَ مَگان الْجیَادِ قهََكَ تم عم بالرياة وَهُو مَْرَوْثٌ, عَيْرَأَنٌَ لاء 
کی د 2 ے۔ح ار دود ٢‏ .ہ7 اث و ہے سال ئا وع الد یی ہوا ی وو و پ 
لايصح على ما هر المَشهون لان محَمٰذدا رم تی يها مع ابي حزیغه کج اة وئي لذا مع أبي يوْسفَ 
ےر 2و 9 


زه کک ,ےئ الہ گی کہ ۔ ود ۔ 2 2ص ا ار گے روگ 3 و وسے ےہےیدے 
ما وَلْفَرقَ لِمُحَمَّد ية أنه فض الزيوت ليستوفي من عينهاء والزياقة لاتمتع الِإسِتيفاءَ رَد ت 


2ے 9 6و ردو 2 9ے سے سے ا رو عو ہے ےد دی ہے 3ے 3 
بالهلاك وض الرَهن توفي من مَل آخَر فلب مِنْ تقض القبْضِ وَقَد امن عِندَۂ بالتضمِيّي. 


ترتجد: او رگا گیا س کہ صت اس میک ےکی فرع نے جب رن خواہ ن ےکھرے درب مکی تک ہکھو ے ام وصول کي اور وه 
صرف ہو کے پچھرا ےکھونے بین کا م وا اود یشور ہے ء علاد٤‏ از میں ال مکل ہر ماقل دا لے کی بناء نیس ہے جج اک بجی 
د ہے اس لیک اس لے میں اما حر ول امام ابوحیضہ ول کے سا ہیں اور ران وا نے لے میس امام اہو رسف وای کے 
مات میں ء اور امام مجر لٹ کے لے رق ا یں ےک رس خواہ ال یکھوے ورا بض کیا ےا کہ ان کے 
یصو ل کر کے اورکھوٹ ہونا وصولیالی سے ما یس ہے اور ہکم کی دج ے استیفا تام ہوگیاء اور رک ہے نای شرو رک ےت کہ 
و ے صو لک کے لپ زا کون ڑ :ا ضروری ہے اوراما م کہ لی کے یہا بھی مر نکوضاصن باکر کون ڑ اکن ے۔ 
الات : 
ڈڈالزیووف کے الجیاد مر ے۔ التضمین 4ضا بنانا۔ 

رہ نکا می تفل ے تزع ؟ 

صانپ پار اے ہی کح حرا یک راۓ بی ےک رین والاستلکوی ستعاں او سی میں سے بلک ےس درن 
کر ےک عاصل ےس ےک ہاگ ری ن ےک یکوسو(٭٭ادرہم جی دصار دیا کرای سےسو(٭٭۱) درم نےکر اپنا ترش وصول 
کرلیا اور ان سو( ۱٠١‏ )ورت عمکوشر کرد یا اورشر کر کے کے بح علوم ہو کرای نے اہن رش کے کوش بن سو (٭٭۱ )درا جع مکولیا 
تقاوہکھ سے یں بک کو کے تھ و اب امام م وی او رابا مہ وی کے بیہاں قرض خواہ انا عق وسو ل کر چک اورمق رش اراک 
رو عرش ہوگیایکن ب ت امام الو لوست وتو کے ہا ں رخا مکو ت س ےکردہ دوسرے وکو ورام مرو شسکو 
دس کراس ےکم رےسو(٭٭۱) درا ہم وصول اکر نے بال ستل ے اورمتلہ رٹ کوای تر )کیا گیا ےکن تفر درس 
ہے اورمتلہ دی نکی طرع متلہ رہ کی “تل اور اکل ہے »کی وک اسل میں امام مھ واو امام انم لی ھی کے مات ہیں ج بک رع 
یس امام ابو لوست ولچ کے سا ہیں »ہیل رہن سیل دین برح ہوتا تو اک کی طرح رہن وا لے کے می بھی اما مہ وید 
ا ام انم وی کے اتید ہے ای شع تفر کی طرف اشار کرت ہے صاحب برای ےکی یہاں قیل سے اسے یا نکیاے۔ 


7 ادا جلر(م) DIOR‏ کت یا ا رین اورکر وی کے اکا م وم ئل ۲ 

والفرق الخ ا کا عاصل ہے س ےک تم بناء ادرف کو درست مان لس تو امام مھ ولیہ کے اصل میں امام ام یھ کے 
اتک اورفرم یل امام او لوسف ایی کے سا ہو ےکی وجے ےک اکل مین دبین دا نے مکل می سکھوٹے درا ہم پر قب ہکا مقر 
ین درام ےت کی وصولیالی ہے اور درا مم کون پان استیطاء سے ما نی ہے کیک ہم پیل عون کہ کے ہی نک ہپھ نس کے 
لیے یہاں جصولیا ی تق ہوسائۓے ےکی اور یرکو کے درا بھمکووصو کر کے چون ر خا ہے یں خر جب ی کروی ہے اس لیے استیفاء 
مز بل نہ ہیا اور اب واا اور مد لون دوفول ایک دوسرے کے جن سے برک اور ہی ر و ہو گے _ 

ال کے برخلاف رن وا لے نے بی مرمون بر بط کر نے سے مر کا مشر ہے ہوتا ‏ ےک ال کی دجہ سے اس کے د نکی 
وصولیإ ی پت اورم کر ہوجاۓ اورری نکی فیادبردودوسرے"ل اور خیرم رون سے اپناد بن وسو ل کر نے اور ہل اکت کی صصورت مل 
جن ٹن نک ا ی ا نک ےی ے وص ولیا ی کرک ہے اس لیے اس ہلاکم تک صورت میں جو استیلا ء ہوا ے ا سے پوڑ 
کر کے فلا جس ا سک تم کا ضمان دا یا جا ےک اور برا عضما نکوم ہو نکی چگ رکھا جات گا کہ اس کے کش مرن راک 
سے اناد بین وسو لکمرگے_ 


ا 9 : 
7 انگسَرٌ ری قفي الوَجْہ اول وھو ما 5 گات فيمتة مغل وزنه عند آپي حییفة ن ۴77 ا 
ود۶ ووو ک گار ے ر دو 


بست ورا : يبر على الفگاك. رنه لا وَج الى اَن يذهب سىء من الینء نه يَصٍیْر قَاضٍیا ديه 
بالْجودة على الإنْفرَادِء ولا الى أن یگ مع النْقصَان لک لہ من الضَرَرِء يره ِن شَاء الگ کا لہ 


ہے بجی ر د ر ث ووو ووت 


و سرت a‏ ن رها عند المرتهن والمكسور للمرتهن 
ا 


بالْمَانء وَعند محمد لی اِنْ 7 ھ7 تاقصًا وان شَاءَ جَعَلَهُ الین اعبار لحَالة ة الانکسارب بحَالَّ 
الك ودا نه لما تَعَدرَ ر الفگاك كذ مَکَانا ضار بمَنزاة یہ رفي الاك الحَقْقِي مَضَمُوَنُ بالدیيٍ 
بالاجُمَا فکذا فِیْمَا هر و في مَعتَا : ۱ 
زچه: اور اگ اوا ٹوٹ جا ۓ او ہی سورت میں (اوردہ ہے ےکہ جب او ےکی ست ال کے وز کے براب مو ) حرا ت 
ین بی ے ھال راہ کو رن بچنٹرانے ےیدرک کیا جا ۓے گا کیرک وی قرش کے سا قط ہو ےک یکو کی ور یں ہے 
ال ےی ےک مجن صرف گی کے ڈرلچہ اپتا قرضہ پانے والا ہوگاء او رصان کے سا اسے ڑا کے کیک یکوکی ور ٹیس ہے 
کوت اس می را نکا ضر ہے لپا جھم نے اسے افقیااردے دیا اگ ر چا ےا ا ےک ہ کوش جرا نے او اکم چا ےت مرک یلوا یکی 
قب تکا ضا بنادے خواوئٹنش سے ہو یا خلاض ئن سے اور تمت مرن کے پا رن د ےکی ء وٹ ا ہوا لٹا نھان اوا ,کر ےکی 
وج سے مرک نکی لک ہوگا۔ 

اور امام یی کے بیہاں اکر راجن چا سے نو نقصا نکی عالت میس لو ےکومچھٹرانے اور اکر چا سے تو اسےقر کا وش 
مراد ے عائنتں اکا رکو الت پل کت تیا کر سے ہوئے ء اور یمم اس وجہ سے ےکہ جب مفت پھٹرانا یز ر ہوگیا تو ٹوا 


اف 2 ۴ 


QELS AREER SBIR مھ‎ liy 
پل اکت کے در ہچ میس ہ وکیا اور شی پل اک کی سورت میں عون قرف کے بد نے بالا ماع کون ہوتا سے اپا اس سورت یں‎ 
بھی مہو ن س ےک مون موا جو ہل اکت کے مع میس ہہو۔‎ 
اللغاث:‎ 

ازس ر و2 الإبریق لوا الفکاك ) رار ۔ وإیفتکہ 4 پارو اے۔ 


ران س رکھا لوٹ ٹوٹ جات فو ا کم : 


ال سے لے جو بک گی وہ مرون لو لے کے پلاک نے کی صصورت ی ی اراچ بت ے وہ اس کے لو کے 
ے تاق سے جس س کا اکل یہ ےک اگ رمجن کے پاس مرون لٹا بلاک تہ ہو پللیٹوٹ جاۓ اورا یکی وچ ے اک مالبت مل 
کی ؟ جاۓ کیاکی ہاے؟ ۱ 

فرماتے ہی کاس صورت مال میں می کل میس شن جب لو ےکی تمت اس کے ون کے بابر موو رات ن متا 
کے بیہاں راک یکو رہ سی ٹون ہو لٹا پرا پروی سکیا ا 7ت یہاں را ڑا ےک ووی ی کلیں ڑں اور وولوں ی 
ال ہیں: ) 

O‏ کی کل ہے س ےک را ٹوٹ موا لوٹ وائں نے نے اورٹھ ےکی وچ سے جواس ینف پرا موا ےا یکی وج سے 
درن یں سے تین درب مک مکمردے اور اس عصورت ٹیس ھن کا صان سے بیکش جودت اورا خت سک یآ ہے ےا 
کے اص رین و سے جن دب مک کرو ہے گے اور ود تک ھی سے مر نکوین د رکم وصو کر نے والاغارگیا چادہا ےءمالاک جر 
اس اموا ر بو شں جود کول اتپا ریس ہوتا اس لیے بیصورت ال سے 

0 دوس ری صورت ہے کرد شش 8 چ ڑکا سقوط تہ واو ر را کن اپنا مو ب لوا وائیں نےکر کو ا کاو ران 
اورد رن اوا کرد ےکن سورت کی باعل ہے اس لی ےک اس صورت میس راک کل موا ضر ےک ای نے ی وسا راوتا رک 
رکھا اورا ے عیب دارلوٹا واج ںی ر پا ےء ای لیے مورت کی بام نے کا راست تالا اورا کورواتڑں بل ے 
ای ککاانقیاردیا۔ ) 

O‏ اہروہ چا ےو مر نکوا یکا ار درن اوا مک کےٹو ٹا ہوالوٹا وای نے نے اورخسارہ برداش کر نے ۔ 

O‏ اور ار چا ےو مر نکوم رمون کی ٹو سے ہو ےلوٹ ےکی تھ کا ا یک ینس ]نی ورام سے پا اس کے غلا جن س میتی 
دنانیرسے ضا بنائۓ اور پچ عما نکیا مق اوران کے پاک رہن رد دے بد مل حب وہ عم کا درن ادا ہک ے فو موجن اے 
مرکورہ تت جو کی ضبان اس کے پاک مر ہوان سے واج کرد ے٢‏ اود جب مرن لو کے ہو سے لد ےکا ضا مو جات ےگا تو لوٹ ہی 
کی لیت میس شائل اور وال ہو چا ےگا۔ 

وعند محمد رز الخ فرماے ہی ںک صو رت متلہیش امام وی کے ہہاں ی راہ لوو واخ رلا کے _ 

O‏ پہلا تیا رتو بی ےک اک وہ مار برداش کر ےلو ٹا وا لوٹا ول نے نے او رع نکو اس کے وی نکی ورام دےدے۔ 


و SSG r ai‏ جیب رن کرد کے اما وک چا 

0 دو ا اقتاد ہے سے ےگا کہ ران ٹو لے ہے لو کو ہی دی ن کا بد ل تر ار دے دے اور حالت اکسا رکو عالت پل اکت تر 
تیا کر کے عون کے قر ضہ سے برام کیا اعلا نکر د ے» کوت جب پہہا ل لو ے ہو ۓ لوٹ ےکی وایکی اور عدم وای راہن اور 
مین کے نتدان کے !کک نہیں سآ اسے مفت ٹیل پپھٹرانا بھی درست کل سے کوک اس صورت می بھی راہ یکا ضر ہے ای 
لیے تر او رح وت چیہ بی 2 رواب ان لوک کے در ے میں شا رک نے اور طرح مرہون لونا لاک ہو نے 
سے و ہد ین سے برک الذ مہ ہو جات ہے ای ط رع لوم ل وانۓ ےک وہ ون سے برک الذ مہ ٣‏ وجا ۓگا رائ اور م٤‏ کا حاب 
ایک دوسرے سےصاف اور ے پاک ہو جا ےگا۔ 


ووو دک ٤د‏ ےئ ہےر ووا Td‏ دور ر 


قا الاسْيفَاءُ عن الال بالمَالَة وَطریقة ان ب يكونَ مضمونا بالقَيمَة ثم تفع الَقَاصَة وَفِي جَعْله له بالدینِ 


و وس شر 


اغلاق الرهن وهر حم جاهلي فان التضهين بالْقیْمَة أو ولى. 
ر چھه: ہم جواب دی کک ہل اکت کے وقت مالیت سے استیفاء ہوا ادرا کا طر یت یہ ہ ےکم رون مون پلقیمت ہوتا 
سے یھر متا ص ہوا سے ج بکرم ہوا نکود ری نکا عون تر ارد ہی یل رک کا اغلاق ہے اور یز اہ جاہلی تم کے اس لے مرک نکو 
قب تک ضا بتانا ی اول ے۔ 
اام کہ بای کی دی کا جواپ: 

صاحب پرایے یہاں سے اما مہ وی کے نظ ری کی ت دی رک تے ہو فرماتے ہی ںکہ بعا آ پک کو رلو ےک وملوک پر 
ت ںکر کے اسے د ب کا قر ارد بنا درس تکیں ہے ؛کیونکہم ہون کے ہلاگ ہو ےکی صصورت میس دی نکی وصول یی ا کی مالیت 
ول تن ےء اور یالت سے وصولیا یکا ریت یہ ےک ھن ہلوک مہو نکی تم تک ضا ن وا ےاوراں تمت 
مقاصہ ہوتا ہے کی اسے پھر سے مرن بی کے پاس رکھا جا تا ہے پھر جب درا ہکن مرن کا د ادا ءکرتا سے فو کن رمو نکی 
تست اس کے جوا لن ےکرتا ہے او رمعا لح ہو چاتا ے۔ 

اس کے برخلاف رہ نکو قب تکا ضا کک بنا ے ای رکو رم ہو نکودی کا عو قر ارو سے یش را نکا الات اورصفایا ے اور 
مرن کے لیے اعتبا ہک یکا ابات ےکم رہون اس کے پا کی موجود ہے اورا کی ہل اکت کے بخیردد ھک نکی کیت میس راق ہو 

را ہے عالانکہ اعتا کی رن اور اغلا رن ز مان جا ہلی تکاط ریت تھا سے شر اح مھ بی نے صاحب شر لت حطر ت مرن کی ز انی 

”لایغلق الرھن“ کے ران سے وخ غ اور دودگردیا سے ال لیے سورت ستل یس ھن 7 جت ان واج سے نو 
ار ۂکاریں ہے۔ 


ےےل س ےبڈ 


رفي اوج الَالِثِ وهو ما ذا گانت قيمته أقل من وزنه تَمَازیة يضمن فَيمَتة جَبْ جَيْدًا مِنْ حلاف جم او ردي 


9 ا 


مر نْ جنوه ونون رتا عندَهء وَهْدًا الاتقا آنا ندحا قکاهر رگذلك عند مکو بل ء لانة بعتبر 
َال انکر بحالة اللاك َلك عند ایم 


7 00 جلرزم) A DDE (OX‏ مس وہنا 
تزجه: او تسرکی صورت می اود وہ ہے سب ہک جب لوٹ ےکی تمت اس کے وزن ےکم سکن آ کے درم موت مرن خلا فجن 
سے مرو نکی دم ت کا ادر سے روک تج تکا ضا ل ہوگا اذر وہ تمت ای کے پک رک وگ ء اور کم تن علیہ ے 
حرا یتین کے یہاں ت ظاہر ےہ ایی امام وھ کے بی ہا “ی س یوک وہ الات اکسا رکوعالت جلاک پر تا کر کے ہیں 

ادر ایا مہ وٹ کے ییہاں پلاکہ مون پالشیمت مون ے۔ ٠‏ 
ت ری مور تک وضاحت: 

صاحپ پرا ے نے وج غا یکو بیا نک نے سے بحل جال کو ای لیے میا نکیا ےک وج عا سیل زی رہ ےء اس لیے 
انھوں ے٦‏ پ کے ددائی ومک کا کر ےکی غل سے وجال فکووجائی سے بے یا نکی ے یسیل ہہ ےک اراو ے 
ٍ2 0 ےم موی لو ٹ ےکا وزان تو دس درہم ہوئیکن ا کی تھ تآشھ در ہم واو ای صورت میں حط زاین 
ےتا اورترت اما مہ ول سب کے بیہاں ر٤‏ نکو قب تکا ضا بنا کرای تم کو سی کے پاک رن رکھا جات ےگاء چنا ا ا 
رمو نکی ضلا فل سے عمان دیا ہے اسے جید مال د بنا ہوگاہاں اگرمرمو نک یجن شلا درا می سے ان د ےگا راس ے 
ھٹا اور رڈ کی درا م سے مان دبا واجب ہے اک سودادرر بالا زم نہآۓ- 

وھذا بالاتفاق الخ فراتے ہی ںکہ اس صورت مم ںبھی مرن پان پلقیمت کا وجوب ول وم حرا کین ےہا کے 
ہا ںا جھ یس٦٢‏ ہے ال ل کان کے ییہاں ہی صورت می ںبھی مرو نکی بلاککت مرن بیان پالقیمت ہی واج بکیاگیا 
ےک ابا مھ وو کے بیہا کی اس سورت نیل مان بالشیمت کا دجو ب کک سے ب ے سے کیہ ی صورت می او بی قورت 
سےاکھوں نے م رمو ن لر مون بالعد ین راردیا تھا 

a 0‏ کے یہاں جضان اتی کم ےوہ 
ال وج سے کہ وہ عالت اکسا رکو عالت لات تیا کر کے مہو کو مون ا کن کک وک ٹک تمت کے 
برای ہوتب و ومون بالد بن موا ےجیک لی صورت میں سے اور جب مہو نکی تمت دی نکی تمت سے اورد بن ےک مو 
ےلو وو مون ای ہو e‏ جگ م مو نکی شر ت اوو رق ےک رش ی سے ای لیے م رمو مون 
پالقیمت ہہوگا۔ 


فى وَج الثاني وَهُوَمَا إِذًا بُ ت فَيمَتة ار من وزنه انی عَشَر عند آبي خَييْقَة و سم 
9 9 000.7 روو 
قَیْمَيه وَنَكونُ رَهُتا عنده» لان ابره لزن عندة رة وَالردَائةء قان گان بغار راورن 
و ۶و 2و ر 

ْمَل كله مَسْمُوْن ون گان بعْصْة قَبعْضةء وَهدذَا رى الْجَردَة ابع لِلذَاتِء وَکَلی صَار الأضل تَضُْرْ 


وسر او 


استخال ان یَكُونَ التابع مان 


تنجد: اور دو سورت مُل اور وہ بد ےک جب لوٹ کیا بت اں کے وزن سے زیادہ موم ارہ وم مونو امام اإوطیز 


ا کے یہاں مرن لو ےکی ری تم تکا ضا ہوگا اقرف رع کے پاس ران موی کیہ (ا وای ریو بے می ابام 
صاحب بھی کے بیہاں وز کا اقتبار ے کہ جودت اور روا۶ تم کا * چناج اگمروزن کے اتپا سے پرا رمو مون ہو پور کو 
تمت کے اتبا ر سے شمو ن قر ار وی جا ےگااوراگ رض مہو مون موتو کو( ہی جیے شی )شمو ق رار دی جا ےگا اور ے 
ماک دجرے ہ ےک جودت ذات کے تاف ہے اور جب اسل شون ہوئی تو جائع کا امانت موتا ھال ے۔ 


دور ی صور کا يان اور ایام صا ح بک راۓے: 

ا مپارت کا ےکی دوس ری حالل کا پاك ےک کل یہ ےک ہاگ رلو ٹ ےکی تت اس کے ون سے بادہ تر 
شلا لوٹ وس درت مکا ہواور ا یکی تمت بارہ درم موقو اس صورت میں حرا ت فقا ے احناف لاف اقوال ہیں چنا ابام م 
وٹ کے ییہاں مرن پور ےلوٹ ےکی قب ت کا ضاسن ہوگا اور وہ تست اس کے پاس ران وی ء اور جب را جن ھن نک قر ض اداء 
کر ےگا نو اسے وہ درا میں گے ء ای لی ہک امام صاحب اوہ ا مدال ر بے ٹیل وز کو اکل ہا کے خی اور جورت اور رواک 
ان 2 ہا ںکوئی انبا ریس ہے اب اکر وز کے اظتہار سے لرا رمو مون پوش مرو یکا وژن د کے عم وزن مونو ال 
مورت میں ورام رہون ھن حیث ری ون ہوگاء او راگ رین مر مون من جیٹ الوز مون ہو پاش طو رکم یہو کا وزان وین کے 
ون سے زائد موتو ا صورت میں قب تک کی :ت <صہ ہی ضمون ہوگااور شی امانت موک( عنا ا ہام )ہیرگ یمام صاحب ولچ کی 
ال اور وچو ب مان کےسللے میس ا نک بڈیادکی پاٹ سے اوراس اکل کے ٹیش نت ر صو رر مسن بیس م مون چوک با تتلا روزن ورا 
کون ہے اس لیے اس پور ےکی تس تک مان داجب موگااور وہ وز ن پارہ ددم سے ال اھمتکن پر بارہ در کا ضمان واجب ہوگا۔ 

وھذا الخ فرماے ہی کہ امام صاحب 25 و کے یہاں جودت ویر کاکوٹی اتتا یں ہے »یوت جودت عو اورا سے 
اوروزان اکل اور زات ے اور جب اکل مون ہو پچ رعش او رتا بھی مون ہوتا ےہ ورنہ اصل اورا ےکم میس اختاف 
ہوگا ملاک دوفو ں کا م ایک ہوا سے اورصورت لے شل چوکہ پود سے مہو ن کا مان اجب ہوا ے ال لیے مرن بر وزان کے 
اخقپار ے مر مو نکی لپارئی تم تکاضمائن واجب ہوگا اور مون کے کی کی جز واو وجو بان سے ی یں قر ارد جات ےگا۔ 


وعند أبي وس جن و ا اسداس تیه زکرم 0 سداس ابرق 1 بالضْمَان 
ووو وڈ 7 مم تھا وو پ0 مشش 
a‏ حَمْسَةٌ اسداس الْمَکسُور ر قعندہ تعبر 


الجودَة اجس ہس دو EE‏ وھد 2 لع مز 
ڈیا لی تر عة قبل خاي جنها وهي تَر ار ورن گا لا مر : عند الْمُقَابلَ 
سر سو ہس کک دس ے و ج5 وود 


بجنيها سَمْعا فا اعَارهَاء وَفِي بيان ل محم للا نوع طول يعرف في مَوْضوه بن الوط 


ت ۶ 


وَالزَيَادٌ دات مع جُمیع شعبها. 
کیا : اورامامابوبیسف وی کے یہاں مجن لوٹ ےکی تمت کے سے کا ضا کن ہوک اوران اوا ہک ےکی و سے لو نے 


2 آ ال چلر ۷۳ EEE DIES‏ رشن اورگروگی کے اجام ونای 4 
کا چ مان کا ہوگا اور اکا سمدیں سے ال ککرلیا ہاے گا اک رہن شاع نہ باق رسے اور رسس لو کے ہے لو لے 
کی چ٠‏ کے سا تد رہن ہوگاء چنا امام ابدایسٹف ول کے یہاں جودت اور روا کا اتپا رک گیا ے اور تمس کی ز یوی کر وز نکی 
زد ےکی سہےگو ککرلد کے کاوزن ی پارود ہے اور ماس وج سے ےک جورت بر ات خودضقوم ے بیہا تک 
ک خلا فی ی سے متنا بل کے وقت ا کا اخقبار موتا ے اور رلیٹش کے تصرف می اعتبارہوتا ے الہ چا یکس سے متا ب لہ کے وقت 
ا شرل تک دجرے جود تکا اتانس ہو لپا جوو کا انبا کر اکن ہے_ 

اور امام مم بای کا تو ای ییہاں میا نک نے ٹیل پحوطواات ہے سے اس کے متنا م ی سوم اور ادات ٹیس ال سک تام 
شماخوںسمیت چانا جا سکیا ے_ 
اللات: 

اسداس مز کی تن ء کے یف رز 4 کر ہ ہوناء ہدا ہدنا۔ پل متقو مہہ قابل تمت 
دوسرکی وج ےتا امام اورسف افو کاتول: 

اس عہارت میں وہای کے مل امام بیس وڈ اورا ئگ ول کے اقوا لک ہیا نکیا کیا ےہ امام ابوبیسف تی 
فرماتے ہی ںکہ جولوٹا و گیا ہے اس کےکل و صے کے جا ہیں اوران یش سے پا و ںکی قب کا مرن سے تما نمیا جائۓ 
ادرماہر ےک جب مرن پا صو ںکاعمان دے د ےک تو وہ پا ےا کی اتی عبت ل شار ہوں گے اورا نکی تمت بر سے 
گے پا ران ہوگیءاسی رخ بای صو ںکی ثبت کے تیراو لے کے چ وتصوں میں سے جو ایک حص تیا سے وو مرن کے 
پا دکھا جا گا اک شید د لاڈ مآ ئے کیک شیوع رین کے لے تال اور نر ال ہے رمال یام المت وی نے 
جودت اور ردام تکا اختبا رگیا یا سے اور ای اپار وچہے تہ تی زی دف کووز نکی یادل ےل قراددیاے اور پر ےوز نلو 
ارهد رتم شا کیا ہے ای لیے لے کے چ ع کے کے ہیں۔ ٘ 

وھذا الخ صاحب پرابیفرماتے ہی ںنکہامام ابو رسف وای ے جو روات اور جود تکا اتا رکیا ے ا سکیا دج یے سے کہ 
جودت بزات خودنقوم ے او اکر خلا کاش سے ا کا مقا بل ہکیاجاۓ شلا عد م پا ندکی کے متنا ی سونا مونو پھر ا نی کی جود تکا 
اغبارہوگ اوری سے تبت نیا جات ےکی ای طز ںا سی مرش نے ہوا مرش سوت درا مکوسو(*ہ۱) ری ورام ےوش 
دی ےک صرف جیر ےتا ال سے افد موی > کوت مریش کے تصرف میس بھی جورت اور روا مم کا ابا رک گی یا سے ان 
فو یرول سے ہے باتک کر اسک کہ جودت پات شود شقوم ہے اور خلاف یس سے مقاب کے وتک اس ےترم ا 
اود ادا ہرہوگاء الہ بی مم کے مہا تھے تا سی ےکی صصورت بی چوک شرت نے یی جود کا اختبارکرنے سے ککردیا ہے اس 
کے نے بھی کی ساد کی ہے کر چولگ خلا ٹس سے مقا بل ہکی صورت میس جود کا اختبارکر نے کو گی عمانحع نیس سے اس 
لیران کے باب میں ہم نے ا کا اقب رکا ےتا کرای نکونقصان سے بھایا چا کے_ 
صاحب بنا ےک تایا ہوا ط ربت : 

صورت ستل یں امام ابو لوست رای نے مر نکوجولوٹے کے پا ریم صو کا ضام کہ ا یکی E‏ 


9 8001 جلرم) ہر ضس یہ۸ رشن اورگروئی کے اکا وس ال جا 
اک وزا نج یکردیا ے صاب لاب ے ا ںکا ر یقہ ہے یا نکیا ےکر لو ےک دزن دی درم مو یسا کیہ انس کل میں ےو 
کن ن نت ان وی نک ہگ روواورد یکا دس ایک ورتم اور ایی درب مکا دول ہوں گےء اپ دزن س جب مقار کی 
و لو ےکاوژن ا درس سآ ٹھ درم اور ایک تیا ورم روگیا اور چم نے لے وی درم وزان مکل کدی ماناے 
الا زی طور پرلو ےکا سے چہ بنا پا دس درم ہوگا اوران دی کے سات ایک سد جوا نک درکھاگیا یاد ھی وزان کے سات لابا 
جا گا اس لیے ال جوانے سے ا کا وز ن بارہ د رکم ہو جات ےگا۔ (بتاہہاا/ ۷۱٦‏ وزان العاے) 

وفی بیان الخ فرباتے ہی ںکہ ترت تہ لی ھی نے اس لے بر ھی نماصی محن کی ے اور ٢۹‏ اصلوں ت لک کے اسے 
وضاحت کے سا تج ایا سے اس لے مزیتخحیل کے وط اور زیادا کا مطالع گر سی و سے بنا جلراا ل٦٦٦‏ سے کر 
ص۹۱۸ کک می بھی ا کی تھلکیاں موجودہیں- 
قال ومن باع عدا على أن رهه المشْتَیْ َا بيه جا اِسِْحَسَانًء وَالْاسُ ان لَاَجُورَّہ وَعَلی هدا 


و رس و ور ھ سے ے سو سر ٤و‏ وھ عو سے د و وھ نے رر کے و ہے سے اھ کے بی 
القياس والاستحسّان اذا باع شیئا على ان يعطيه كفيلا معَينا حَاضرا في المجلس فقبلء وجه القیاس انه 


ہس ر a:‏ 


ر ق2 E A‏ ۾ ردو ہی مرو یر و کرو سر3 2ر9 ص ا دھٴ ود و روہ 
صفقه في صفق وهو منهى عنهء ولانه شرط لايقتضيه العقد وفیه منفعة لاحدهما ومثله يفسد الب 


ج بیع رجه 
اسان أله شَرْط ملانم فی ن الكفالة ارهن للاسييقاق أله يانم الوَجُوْبَ. 
ترنتجد: اور تی شش نے ای شرط پر فلا مکوفروض تک کشت ری اس کے پا کون ھن رین ر ےک ت اھات ے ہا سے 
لن تیا ی ىر کہ چائز نہ مو اور اک تیا اور اتان بر پمورت ےکک نے ال شرا اون چزفر وض تک کشت ری اح 
کوکوئ یی نیل و ےگا چوک میں ہواورو انیل پالم تکوقبو لکر ہے تیا ی کی دیل ہے س کہ ہے صفقہ درصفققہ سے الاک ال سے 
مت کیا کیا ہے اورال ےک کہ ہے ایی ش رط ے جوخقتناۓ عقر کےخلاف ہے اوراس بل اق ین ٹیش سے کی ای یکا بھی سے 
اورا ی طر کیش رط ئ کاس دک درت ے۔ 
اتسا نکی د کل ہی ےکہ بش رط عقر کی کے مناسب ‏ کوت کنا اور رہ یوی کے لیے ہو تے میں اور تیان وجب 
رک ےر 
اللغاث: 
طاصففڈ شی معا مہ عقد۔ إلایقتضیه عق اک تا ضا رع _ و متفعة ) فا تہ ڑم لئ م متاس ب موان _ 
جم بش رط ار : 
ورت مت یہ ےک ہاگ رکو ین دوسرے کے ہا تح اس شرط بے فلا مکوفروش تک ےکیتمارے پاس جومو ای جو _ 
تم میرے پاک رن رکودواور چب ر ادا کرو گے انا موی وائں لے ینای ال ش رط کے تھ جاک ابا خلا خر وخ تک ےک 
لس عوقد میں مشت ر ی کول ا و ن ال 
ان دوٹوں سورت ں یس حضرارت فقہا گرام کے یہاں انرک اختلاف E‏ اور عقر جات ےکن قبا ےکرام کے علادہ رو 


7 ال جلررم) AREER BRIER‏ رین او کرد کے امام ول چا 
غو ںکا اس میس اختلاف ہے ان مٹش سے ایک قاس سے اور دو سر ےکی صاح ب کان م خسان سے چنا اا وک ہا ۶ے 
تیا کی وکل ہے ےک جب یہاں دشرا کا محال مور ا ہے نے اس بی رہ نکوداخ کر ےک یمیا ضرورت سے بیلصفقہ نی 
صفقہ ےی ایک عقد کے انر رورا عت کنا ے مالائ یں صفقة فی صفقة سے کیاگیا ہے اس لیے اس جوانے سے قا سے 
تع جائزئیل ےہ تیا سک دوسری دیل ىہ ےکہ رش تتا سے عق کےخلاف سے بائ ںیک اکر با رش رط نہ لگائے فو ازر سے 
عتر ت تر ی لول چ رک رکنا ضروری کی ے اور پچھرا سس میں باقع کا تھے سس کی ان شر کی وجرے عق چا یں کات 
وجہ الاستحسان الخ فراتے ہی کم نے صور ت ستل یا کو ر کک کے ا خساا کا دن تام ا ے او رق کو جار 
قراردیا ہے اوررئئن رک اتیل بنا ےکی شر اگرتفناے عقر کے موان کش ےا اس کے تال فک یں ہےء بک ا کہا او یری 
کے ات فو رکیا ہاسے تز شرطخقتضاۓ مقار کے متا سب بی سے یوگ فلا مکی غ یا ری اورااں بے !حرشت ری پششن واجب موک اور 
رن او رکال سے ای وجو بک میا قور ے۔ اس لیے ان دوفو ں کیش رط لگا نا درست اور چا ےلپ اتر تق کی ار ے۔ 
دا گان اميل حَاضِرًا في المَجلس والراهن معا عتا فيه المَصٰی رَھُو مَلیْ صح المد ودا لم 
انار لع فقس وو گان عاي فَضَرّفی المَجلس وَقبلَ صَحٌ. 
تنجد: ج ل ن و ان انی مونو م نے اس ںیک انبا رکیا سے او رن عقر کے ماسب سے اس 
ق بین اکر رئن اوکقی لین نہ ہوں کٹل نا تب ہو بیہا لت کک عات ین ایک دوسرے سے دا ہو کے ت چہالم کی 
وج ےکفالت اور رئ کے نق با تی نر ہے اذا یں شر لکا اتاد با ر کیا ای لے عق فا سد ہوجا ےگ اور اگ رکیل نا حب تھا بچھر 
ماس میں حاض رہ وکر ای ن ےکفال تکوقیو لکرلی تو عق ہو جا ےگا ۔ 
اللَات: ۱ ٰ 
پآحاضر 4 وجود و[ معین پہشان۔ ملائ ما سب۔ طلافترقا چ4 دودوفوں دا و گن 
مرکورہ لل مر رفیل: : 
صاحپ رای فر ہے ہی ںکہ اش میس جوم نے ا خسان عت ہک ہار قار دیا ے وہ جواز اک صورت یل ے ج بش مرہون 
اش ںیل لس عت ر میں عاضر مواور و ءکفا کرو لک یکر نے لیکن اگرشی مون ن ہو نی لگ 
س موجودنہ ہو پا مو جو وہ وکر دوقیول کر ےت ان صصورتوں می عقد ہا گنی موک کی وک کی کے اندر رک اکنا کی جوش رط کا کی 
سے درتقیقت اس کے دو پپہلو ہیں ء(١)‏ لف لکا اور )٣(‏ مق کا اور لفیا کے اعتپار سے نے وای ہے صفقة فی صفقة ے اور نا جچائز ے 
یی اک قیا کا کی بجی تفاضا سے مان معن کے اتبا ر سے ریش رطاخقتناۓ عقد کے مناسب سے کوت اس ےم یکا ای یور 
ہے اس لیے م نے رک aa‏ کے جائز ہونے اورقیو کر ےکی صصورت میس شرط کس یکا اتب کر کے عمق رکو 


ر AREER DIES Sr ali‏ رن اکر LL‏ 
چا رار دیا سے اور مون کے تین نے ل قرو اول کر کی صورت میں ش رط کے لف کا اتبا رک کے 
عق دک ونا ا قر ارد یا سے ؛کیونکہ اس صورت یں صرف حشرط یش رط رہ چا ےکی اور لفت کے اختبار سے وہ اٹاک لک کے اسے صفقة 
فى صفقة ناڈ ا ےکی اود ظا ہر ےک صفقة فى صفق ةت جات ے اس لیے ا ی ورت می عق ری نا جائز ہوگا۔ 

وو کان غائبا الخ ا کا حاصل ہے الیل بوق ذالمجکش می ماض رکس تیا کان حتعاقر بن سس عقد سے چدا 
ہونے سے لے پیل وہ عار مکی اورا ےکنا ل تمو کرای تو پار سے ہکیونکہ اب ق رلک کن من اعی ا ن قن م وکیا ے اور 
ازروۓے شال بب حرط جات اہی ے۔ ۱ 
زار ام ري ن قلي لن تم هر علیہ ول قر ما ر ر ال إ5 رط في نع 
اة السَشْرُوْة في الرهُن يلرم بلروْیہء وحن قول الرّهْٰ عفد رع مِنْ 
جاب الرَاهنِ على ما نا و جير في الْرّعَاتِء ون الان اجار إن شَاءَ رضي برك الرَهُن وَاِنْ شَاءَ 
سح الم ل وص مَرعُوْب فو وتا َي ال به َير برای ل أن بذع الى امن حا 
حول الصو أوْيَذقع ية ارهن رَه د به اسيا بُ علی الى وهو الْمة. 
تنجد: اوراگرمشت زی مہو کوپ ردک نے ےک ہا کے تو اس بے جرک سکیا جات ۓگاء ابا مز ولف ماتے خی ںک ج کیا جائے 
گا وتک رن جب تن مس روط ہہوگیا فو وہ تقو تی ج بیس سے ای تن ہہوگیا کے دہ وکا لت جو رن شروط ہولپ ذا ی لا زم ہو نے 
گی دجے رہ نبھی شت ری لازم ہو جا ۓگا۔ 

ہم کے ہی ںک رہن را نکی طرف سے عق تر ہے مجی اک ہم جیا نکر کے ہیں اورتبرعات مس ہیں چلناءیلن کو 
اضار ہے امہ چا ےل ترک ران برای ہوجاے اوراکر چا سےا کو کرد ے ؛کیونلہ رہن کے کا وصف م روب ےاور با ای 
ہدش یھی ہوا ےا لاس وف کےفوت ہونے سے با کواغیار گال ےک شت ر یورام د ےد ے( تد تیارس موک )کیرک 
”قصوو م کل ہو چکا سے یا شت زی مر مو نکی تست رک د یر ے > کہوک ض ولیال یکا بجی برخابت وا ےاوروہ( ل ) تمت ے۔ 
اللعات: 

لامتنع هر گگیاہ با زآگیا۔ و[تسلی م سپردکرنءحوال ےکرنا۔ رھ اس پہ جر اور یرک کی ہے کی ۔ 
تر ع زیادلی۔ نفل ) خی واج بکام۔یعخیر 4 بن دکر لے نجن لے۔ الاستیفاء ‏ مایا ۔ 
امام زفر بش کا ا لاف اور ومل: 

مورت ستل ہے س کاک ہا نے رہ نکی شرط کے سات ایتا خلا فروخ کیا اور رہن عق میس سے م وکیا کی جب د ےکا 
وق تآ یا شت ری مہو نکی پروی سے انکارکر نے لگا ہمارے مہا ں شت ر ی باس سل میس جن سکیا ہا ےگا کان امام زفر وی 
کے مہا ترک بج رکیا جا ےگا ءکیوکلہ جب تع می رہن مش روط ہوگیا تو کے کے قو کی ط رر ایک نی وکیا یے اگ سی راجن نے 


[ê 
6۹ 


7 بل جلر(م) ۱ 2 ط SUE‏ کے وروی کے اظام وای 
دورس ےآ و یکووکیل بتاک جب دی نکی اوا سیکا وت تآ ےک وم مرو نکوفر وش تک کے می راخ رہ ادا مکرد ینا تو بی وکات لا زم 
ہوئی اور وکل ن راہ کو وکالات سے معززو لن ںک رککتاء ای طرح صورت ستل یں کی عقر رین کے یں لا زم ہوگا اور اور اکر 
مشت ری م رمو کی سپ ردگی سے اڈکارکرتا ےا ای ےج رکیا جا ۓگا یوک واج بکیا سپ ردکی کے لیے ج رکیا ہا کا سے ۔ 

ونحن نقول الخ صاحب پراے مارک دمل با نکرتے ہوتے فرمات ہی ںکہ بھائی انل میں جیا نکردہ ہمان تنمیلا ت 
ن ای 00ت ہےادر بیضاب ٣م‏ ےک ”لاجبر فی التبر عات“ ی ت رمات یں جرس چتاء 
اں لورت ستل شت ری پر جج کی سکیا جائےگال بالودو ہاتڑں یش سے ای ککااخارہوگ: 

(١)‏ دوبان کے !خی ری یکل کر نے او وت پش یت جک سا 

(r)‏ ۰ .2ضس O TT‏ ن ا کی وجہ سے ادصار ما لکر نے بر رای ہوا تھا 
گر سا وا ےار لبا کو عم لکرنے اور تےکر کا اخا رق ےگا ہی۔ 

ا ںار شر لی مرہون سے انار کے ساتھ کان وا کرد سے یا مرہون کے ہا ا کی تمت رن رکھن جا سے 
ان دونو ں صمورتوں می اگ کا اختیارساقطا ہو جا ےگا یدنگ ہی سورت ی کین اوا رگن ےکی صورت می با رکوس پا تصو رین یش یل 
کا ےے ال لیے رک کا محال راب بے سود سے اور دوس کی صورت ٹیش ا ےم رمو نکی مالیت کل ہے اوریر استیفا وکا موت مالبت تک پے 
ماک ہہوتا ےا لیے اس سورت ںو یا رک یک صو ری کل ےا ای صورت می بھی با لع کا خیارساقط ہو جا ۓگا۔ 
ال وَمَن اشترای وبا بد راهم قال بني نيىك هدا الت ى ااك لمن قالوب رهن ES‏ 
بما ينب عَنْ مَعْتى الرَّهُن وَهُوالْحَبْس لی وت الاغطاء موی کہ نعي تی ماب الْكفَالَة 
برط بَرَائّة الصُلِ خَوَالة وَالَْوَالَة فِي ضِةٍ ذلك کَفالہ وقال زقر زا ا ايكون رھتاء ومغ عن آبي 
سف 7 یمم ارهن ويحتمل الإيْدَاغء وَاعاني الما فی برت , ناف 

مالا قال اميه بيك أو مَالِكَء رنه لگا قَابله بالدَيْن ققد عَينَ جهة الرَّهْيء فلا لما مده إلى الإعُطاء 


3 د‎ r 


عَلم أن ماده الرَهُن. 
تنجد :اھ مکی نے ا ا ا کک سکیٹراخ بیدااور بح س کہا م ا کچ ےکو کے لو 
ھال ت کر مل یں ن دے دوں یڑ ارک موک کیو شت ری نے ای جم ادا ءکیاے کی رہ یکی نہر وتا ے اور وشن سے 
کے وق ت کک کڑس ےکور کا تا ےاورکتو وی معالٰی بی کا اختبار وتا ےکی کہ براضمت اکل کیش رط کے ات ھکال حوال ہو جاتا ے اور 
ا لکد میں والکفالت ے۔ 
امام زفر ون ولچ را ے ہی کہ وہ پٹرا رم نکیل ہوگا اور امام ابو لوف ھی ےکی ای رح مروگ سے کوت مش ری ک 
مك کہنا رک نکا کی اال رکتاے اور ادا کا کی اور ایداع دونوں میں اخف سے برا ای کے شمو تکا فیصل کیا ہا ۓگاء 
برخلاف ال صورت کے ج بشت ری نے امسکہ بدینك او بمال کہا ہو یرتک جب اس ن ےکیٹ ےلو د کا متام لشم رای تو 


7 بل جلر(ڑم) DIOR‏ ںای رن اورگروٹی کے اکا وم سال چا 
رک نکی جب تلو شی نکردیا- 

بحم کے ہی ںکہ جب ای نے امیا کفکواعطا تک ورا کیا تو معلوم وگ یاکرر٠کن‏ بی ا یکی مراد ے۔ 
اللَات: ) 
اسك 4 روک نے یہی را ہے الإاعطاء پچ د یناف را ا مکرنا۔ الع رة اختبا۔ اعقو د معاملات- 
ال ویدا ع ابت روات 
رک نکی ایک صورت یل امام زفر الو اوسف چوا کا اتا ف: 

صورت ستل ہے س ےک ای یس نے ےکی ڑا یدااود با کو نیس دباءبللہ ےہ کہ ج ب کک می نتھہارائن تددے دوں 
ال ونت تک بے راسپ پاک د کے ہو2 اب ہواردے بیہاں دہکپٹراران ہوگا جن بک ابام اب پیسف واو کے یہاں وہ امامت ہوگاء 
اک سے کے رین ہونے پہ مار وکل یہ ہ کاک چ شت زی کےکلام سے بظاہ رر کا تق نیس ہور ا ےک کن کے اخقبار 
.10 ر ا سے بای یک شت کی نے أمسكه حتی أعطيك ال کین ریت نف ا کی ورو رک 
کے س کہا سے اور رن می بھی مکی ہونا ‏ ےکہقرضددینے تک ھ رون مجن کے پاک د تا ہے؛ اس لیے اس جوا نے سے ورت 
متلہمیش داور ھک رابا ی کے پا کی رن ہوگا ؛کی ون مع اس میس رہ کا مو جود سے اورکق دیس موا فی یک اتبا ر ہوتا سے 

ا ںکوآپ ای شال ےکی کے کے ہی سک کالہ فول ر سیل اویل وونوں ے6 طا کرک چیا 
جوا لے بیس انیل ری ال مہ موم ا ے اورصرف توا لتو ل کر نے وا نے سے مطالہہ وت ے٠‏ یکن 1گ ہکن ل یش اصل کے برک ہونے 
کی شرط کدی جاۓ پیل ستل یس پا حوالہ ٹیل اس کے برک نہ ہو ےکی شر لگا دک جا نود ہکذالہ بن جات ےگا کیہ براحت اور 
عم برای فک شرط لگانے سے توالیراو رفا لن کے اختبار سے برل جات ہں اور العبرة للعقود فی المعانی 78 
عقر ہو نے والا کال والہ اور جوا کغالمہ بن جات گا ای ط رح صو رہ مئل یں ی مع کے افبار سے عقر رہ ن ہو جا ۓگ گا۔ 

اام زف رج اورامام ابو لیف ول کی رمل بی کشت ری کول أمسك هذا الثوب ٹل ٹیس رک بھی اخال ےاور 
0 ظط و 
ال لورت ستل یل م نے ارک ا کوددی کی طرف کیرد یا ہکیونکہ ولت رہن سے اخف اورک موی ہے ای لی کرای 
کا مان واج ب کی موتا ج بک رکون ہوتا ے_ 

بخلاف ما إذا قال الخ ا یکا ماگل ہہ ےک اگرشترکی نے امسکہ بدینك یا بمال ك کہا ال صصورت یل امام زفر 
وچ رہ کے ا ای ا > کوک ج بش رک نے بدينك یا بمال ك کہا تو گوی ای نے و کا دن اور 
ال سے مقاب دک کے رن کےا ھا لکول یت دے دک ؛اس لیے اب اس سے ا۶ا کی کو کیت یں ے۔ 

قلنا الخ صاحب پرایے پیل کے یس امام زفر ٹڈ اورامام ابو لوست بای کی بیا کر دہ وسل کا جواب د نے ہوئے فرماتے 
ی یکو ہا کی رم کا اتال ران سے یوگ جب شت ری نے اس اک فو بک مدت اعطا ےی یا نکر دک چا راہ رہوگیاکہ 
ا کا متصدرئن ہی ہے ودج ت یں ے۔ 


7 ہے جلر(م) 2 ھا ںی کے رین او کروی کےا ام وای 


ٌ 54 


ا رگن اور ا مور رشن کے یان ل کے ا سے رین داصرءراابی واعداور من داعدو یا نگیاگیا ا 
اواب اک ل مس رین رائن یھنن یش سے کی ایک کے تحر داو رڈ ئل ہو س ےک جیا نکیا جات ےگا ادر ظا ہر سک اعد این بے 
متم کی ہوتا ہے ای لیے بیان واحد کے بع تخر ہو میا نکیا جار با ے-(عای ۱) 


سرس 5ث رپ سر راص 0 


راح ِنَهُمَا اکا اذا ف الذين على قَيْمَيِهِمَاء وها لان الرهن محبزس بک الین کر و کا 
بل جڙي من اَجرائه مَُالقَةفِي حَمْله على قضَاء الین وَصَارَ گالب 
تنجد: جس ننس نے ایک پاد ےکوی دو لام رک رکھا اوران ٹیس ے ای کا خص ادا کرد یا تو بای دین اداءکر نے سے پل 
اس کے لیے اغلام کہ ےکاع کی ہے اوران میس سے برای یکا حص وہ ے جو دی ننکوا نکی قبت نی کرنے سے ان 
کے کے می ںآ ے ء اور پم اس دج سے ےک دہ کل درن کون کو ےلپ زاود وین کے ا اء یں سے ہب م کے سکھیویں 
موا جا اکراداۓ دین ٹیل رامک نکوأپوار نے برمبالقہ عاصل ہواور ایا وکیا بے ہا کے مقر می لن کا ہونا۔ 
اللغاث: 
طاقطسی )اد اکر د ا _ احص مقررہ ہاو وإ ماح طہ ‏ جو اس کے ساتھ تاس ے۔ لاق ی مکی جائے۔ 

دوچ زم رن رک ےک صورت : 

صورت لہ یہ ےک ہاگ ر گنس پد وسر ےکا دو جزار(٢٢۰٣)‏ روپ ترش تھا اور مد نون نے فرب ےی تن تو ےک 
ان نہ ان ےا نیت ات ئک حا تی نے لات لت کات 
و یھ مترو نے فرش نوا کو ای فلا مکی تمت خلا تیروسو(۰٭۱۳) رو ے اوا مکرد ےا گیا اب وہ ال تمت 
0 و rd‏ سے پاکیں؟ ۱ 

فرمات ہی ںکہراجن اور قرو کو پرا قر ض ادا کر نے سے مم کی کی خلا مکووائیں لک کان ے ہاں جب وہ قرش 


ےر ھو رو ی ور ہے رات وی عارے رج ر ے ھی 
احَدِھعا لم يکن له ان بَقَصِيَه ختی يوي بَا ايء وَحصَة کل 


تس کی 
فيب لایع 


) ابا جلر(م) 6 یر BSE EDE‏ ® و رشن اورک وٹی کے اکا ومسائل جا 


کی پر م شن دو پار )٣١١‏ اوا کرد ےگا اپنے دوٰوں فلمو ںکوواپش لک ےکا دارہوگاءکیونہ رہن نشی دوٰوں غلام پور کے 
دن ی بور ے دو جار )٥۰۰۶(‏ روپے کے کو کھیوں ہیں لپا ہے د کے بء کک موک اور جب تک دی یکا ایک 
دہ گی با رگا ال وق ت تک رائ نکوم تن ی رش خواہ سے اسےۓ مرمون س اھ کاک کے کی ہہوگاء کے کی میں ہوم 
ہ ےہاگ ری نے دو رر )٥٠٢(‏ کےگوشس ددا خر یران شس سے ایک غلم کی بہت شاا تیرو سو )۱٣ ١١‏ رو ےمشتر یکورے 
دت اس کے لیے ما ی نشین ادا مک نے سے چیہ بھی لامک ینای کا ملا کنا رس ت نیل سے ای طرع بیہا ںی پورا ون 
اداءگر نے سے پ ھی بھی خلا ماو مرک سے وا لوا درس ت یں ہے٤‏ اور اییا ال سل کیا جار ہا ےت کرای اور دای جلد ازجلر 
رش ادا ہک 001۶ نے قرف کی اکر نلم ادا مکردی ےو ماش رتم بھی ادا مک کے قر کے بوچھ سے آ زا 
ہوجاۓ اور اسیۓ لامو ںکوعمئجن کے تے ےآ ز ارکراےے۔ 

وحصة کل واحد الخ ال جز کا ما کی ہے س کہ رہ ر کے گے دوٹوں فلاموں یں سے چ رای کے صه کی شاخ یک 
طریقہ یہ ےکا نکی تمت اراس تس اوقرس پیم کیا جائۓ اورجس کے حے میس شی تآ سے ای کے مطا بی اس کے 


نے میس ترش بھی شا رکیا جا گا۔ 
7 رٹ ۷ ے 3 و ا رید سر سر کا وہ و ا و یک 
سور رو یس یت 


3 


پت میں الاتحاد 7 2 لت تیر مرگ في اھر ا ری انال 
قبل الرّهْنَ في أَحَيممَا جا 

ا و ی ی ر رکھا سے چھے مال کی س 
کروی نے ممسوطدکی رواییت کے مطااِق کیم ہے اور زیادات شل س ےک جب راہن نے مہو نکامصتی کر دہ حصہ اوا مکر دی تو سے 
اس مرمون بز کر ےک ہن ہے او لکی وکل ہے ےک عق ھر ہے اس لیے تہ کے رق ہہونے سے فر قا ہوک کے جع 
مس ےءاورخا ی کی ہے سےکہاتحاد یکو ضر ور یں ہے کیو عقروں ٹس سے ایک دوسرے س شرو یں ہوتا کیا وکا 


اللََات: 
می ) :ام لاہ مقررکیاءبیا نکر دیا۔ اعیان پچ جزمیں۔ مکحد 4 ایک ےھر میں ۔ یتفر ق 4 مدا مرن 
ہے کید ہوا ے۔ 


زین میں رکی چیزو ںکی عو و حیشیت کی نکرج: 


ان 8ے ظط یہ یا نگیاگیا ےک رائ دوج ار کے کو شلا دوغلام رن رک یا اورالں نے دونوں نمااموں سی و اور 


1 ہے جلر(م) کر نے تی کچ رن او رکروکی کے اما وم سالچ 
مو ٹیس سے یکواھی دن کے جج ےکا لی سی سقراردیاتھاء یہہاں یسک س ےک ران اورم رہن اورمت ریش نے ہن دلاو ںکوش رخ 
یی دوجرار کے مو رن رکھا سے ان بی سے ہر ایک کے مج ےکا در “ی کرد کہ چنو وین مس سے ترسو (١۰٭۱۳)‏ روپے 
28 ے اور منوسمات سو( ٭٭ مھ ) روپے کش ہےء اس کے بحرا نے چ وک ]شی تی وسو( ۱۳٣۰۶‏ روہے اوا کروی کیا 
ال تورث می بھی ود چوک من رن لے ؟ 
۱ فرماتے ہی سک اس سلسلے می بسو اور زیادا ت کی روایتوں میں فرقی ےو کی روایت کے مطا شی ا سورت می بھی 
را جن رن نے چو ووا یں کل ا ج پگ ۔زیادات ل راح ےک اکر را٥‏ نے دولوں مر مون ملاموں A‏ 
ایک فلا مکی تمت ادا کرد یت دو اس خلا مم ومرن ے وای لین ےکا تن دارے۔ 
روایں سو کی ول ہے س ےک جب دا جن نے ایک بی دن کے ایک ہی عقد یس دونوں خلا مو ںکو رن رکا ےو اس 
صراحت اور ون کے عتتا بے یں فلمو ںکی وضاحت سے اس عق رکا وڈ م نیس ہوک اورصب سان دہ ایک بی عق دشار ہوگا اور 
جب ایک ار ہوگا تچ را کا عم یی موک کے پودادین ادا کہ نے سے پل راان کے لے فلا مکو وایی لین تو د کار اس غیت سے 
تھے لگا بھی تکل ہوگاء کے اکر کی نے دوہرار کے عو ملا دولام خر بایان ال نے ایک کی فلا م کان ادا ءکیا تو ران اداء 
کرنے سے پیل مت ری کے لیے ایک فلام لگ کا یس جہوگاءاسی طرح صورت مل می بھی پودادمین اداکر نے سے پیل دائجت 
کے کف یں ے۔ ) 
روا ہی زیادا تک E‏ تر ے ہرخلام کے صہ دی نکی ص راح کروی و درتقیقت دوعقلر ہو کے اور 
عقر میس اتا تم وکیا »یوک دوعقروں یس سے ایک دوسرے کے لی ش ٹنیس ہوتاء او راگ ہم اسے ایک بی عق ما می تب ردان 
کی صراح تک کول قادو نی ہیں ہوگا اس لیے ہے دوعق رار ہوں کے اور جب دوعقد ہوں گے لو ظا ہر کان بیس سے من سکا و 
دی جات ۓگا اںی وای کے مطالہ کا ن بہوگاء ان کے دوعق مو ےکی 7 رک ےکراگر دولوں فلاموں کے ن صرت 
یک ی ٹیش رمک ننکوقیو لکرے اور دوسرے میں کر ےلو کی جات ۓ رات نی عقر ہوتا ہرگ ای ںتہو لکرم چا تہ 
ہوا ءال ےکی رایت زیادات ہ یکوت ال ری ے۔ ۱ 


قال فان رَهَنَ عَينا وَاحِدَة عند رَجلینِ بين لکل واجدِ مِنھمَا عليه جَازٌء وَجَھیعھا رهن عند كل واحدِ 
ور ک ET‏ و وم و و رر تق ر کے ت اوو ا عد عھں ردود رگ وروس ع 
منهماء لان الرهن اضيف إلى جميع الین في صفقة وَاحِدق ولاشيوع فيهء وموجبه صيرورتة مجتینا 

ہے و ا ا 0200 سے ور و ا ا TE‏ 
بالڈینء وَھٰذا ممالا يقل الصف بالتجزي فَصَار محبوسا بكل واحد مِنھَمَاء وَهٰذا بخلافِ الهيَة من رجلین 
ووت ووو 3 


م ےا 9 و اه کے ہے سس کے سر تھ۔ تو نے دے ے رد ارس ڈو 
حیث لاتجوز عند ابي حَييفة عليه ء قان تھَائیا فكل واج منهمًا في نوبته كَالْعَدُل في حَقٌ الآخر . 


تھا : رات ہو ںک امقر ےک چ کو دآدمیوں کے پاس اس قرش کے توش رن رکا جو ان دوفو کااس کے ف ے 
ہو ہا چ اور پودکی چان شل سے ہرایگ کے پاس درکن موی کین ایک کی صفقہ می پور شی کی طرف ر نکی اضاف تکی 


9 الہاے جلرم) BEERS DIOR‏ رشن او دی EL‏ 
گئی ہے اوراس میں شمیو نیس ہے اورک کا م دن ےک مرہو نک دل ہونا ہے + ادر ران چچ وں بیس سے سے ج ووی کے 
و فکوقبو کٹ سکرتا ادا مرہون ان جس سے بر ایک کے و موس ہوگاء اور دو دمیو ںکو ےکر سے کےخلاف سے چنا مج امام 
الوصرف لھڈ کے یہاں مہ چا کیل ے۔ 

راکرد قرش خواہوں سے ایا کف ان ای سے ایک کی بای ددسرے کان مل ادل کے ل ہوا 
اللَات: 

طاضاف چ ملسو بکراء نس تکرنا۔ لإصفقة واحدة) ایک سوداء ایک معا طاشیو ع اش راک مبلا 

لإصیرورة) ہو جانا تب لی ہوجانا۔ لڈام جزی نیم ہونا۔ فا تھائیا 4 پاری مقر رک ی نو بة چ ارک ترد وون _ 
ایک رین دو تول کے ما٠‏ 

مورت ستل ہے سک ایی خیش نے ددآدمیوں سے قرش لیا اود اس قرش کے جوف اس نے ان دوفوں کے پا اپناکوئی 
سا مان شاک ہی یا مو انل دظیرہ رین دک دی تی رشن درست اور چا ت سے اور وہ سان دونو ں قرش خواہوں بیس سے ہر ایک کے 
پاک پر ےکا لرا کن ہہوگا ءکیونکہ بیہاں ایک تی معام اور ایک تی عقر کے تت پپورے سا ما نکی طرف رہ وضو بک ر کے اسے 

ر من رکھاگیا سے اور چون ہم ہوئن ایک ہیآ دی شاف نکی کات بے انی نل انی شک کے اون یں سے چن دک ای 
کے گن دولوگ ہی ںیک کیہ تک تحرو موجپ چو ےلین ا اق کے حدد ہونے سے شوج نیس ہوناء اس لیے ورت سیر 
یش میبو ہیں موک اور ارا امان د یں کے کت پوس ہوگا اور جوک و صف سےم مون یں وی یں موی اس لے ا کا اعتباس 
کال اورگل ہوگا اور ہرایک کے لی وج امال اعتباس غات ہہوگا۔ 

وھذا بخلاف الهبة الخ ا6 ماگل ہی سے کہ ےک معاملہ اور ا یکا م رن سےا لگ اور پرا سے چنا نیہ رم نک رر 
اھان کاخ رت ےکی شا ھان کے ات رت کین سے کی وع ےک ای ی تا ای کی اران 
کو ہہک امام کم ول کے یہاں یہ ہبہ جا یں ہے وتک ہہ لیک اود تفت ے :ام ہوتا سےاورایک ی یز بر دو دمیو ںکا ا 
ضا م ہوا ے اورت ی تملیک: اس لیے تعد دا شختقاقی والا ہبہ چا نیل سے یکن تعد دا اتی والا رن جات ے۔ 
فان تھائیا الخ فرماتے ہی ںک اکر مون کے تلق وونوں قرش خواہہوں نے مہابا کر لی اور ہے ٹک رل اکم رہون ایک 
ہفتہ ہارے پا د ےگا اور ایک فت ہار ے پاس نو ہے درست اور چا ے اوران ٹس سے ہر ایک انی پار مم عاد لآ و یکی 
رح موک اور طرں اکم ہو نکی عاد لآ دی کے پاش ہوتا ے کان اسے مرن کے پا ی شا رکیا جا تا ہےە ای طرحع دوصرے 
ٹر ٹاہ کے پاک جب مرہون ہوگا اڈ اسے اک کے ش ریک کے پا بی شا کیا جا ےگا اور اس رح مرہون وولو کا جع برقرار 


بن 
کیہ ا ووو صا ور & م سی پھ 7 ا وو ور و ے 29 
ق چم رہ عند الهلا عر کل راجو ينها ترق 


رم ف 


حصَتَةء اذ الإسيَاءٌ معَيتَجرٌی. 
تنجد: فرماتے ہی ںک فرش خواہوں میس سے ہرایک پر دین شش ے ا سکیا حم مون ہوگا ء یوک ہل اکت کے وقت ان 
یش سے برای اپنے ع ےکوضصو ل کر نے والا ہوگاءاس لی ےک وصولی ایی س ری ہوکتی ے۔ 
رن کے بلاک ہو ےکا ملہ: 

سورت متلہ ہے ےکر موجو و یکی جال ت می نے مہو کو کم اور نیس مانا کیا ےمان اکر مرون جلاک ہو چا نے تو اس 
وت ای 0 اور ووتوں رگ خُواہوں د بی ا اپے ا سے ص دک ضا ہوگا اور اکر وین شلا ایک زار 
(٭٭٭) ہو اور رولوں کے ای ٹیں 3 ا سو( ۵۰۰ ) رو ہے ہو ں تو مرہو نکی ہلا کیت ے دونو کا د ساقط ہو جات ےگ یوگ 
ہلاک کی وج سے ان مل سے ہرایک اینے د ب نکووصو لکر نے والا ہوجا ےگ اور وصصولیا لی مم زی موی ہے اک لے اب دین اور 
ھرہون شی ری ہو ہا ۓےگی۔ 
َل قان عُطى اَعَدُمَُا ديت گان کله رها في تد الحَر ن جَميْع لين رهن في قد کل وَاجد مهما من 
فرق وَعلی هدا حبس المع ادا ّى أَحَد الْمُمْتَرِيیْنِ جِضَتَة من امن . 
تتجد: فرماتے ہی ںک اکر راہن نے ان ٹل ےک ای یکا دین ادا مکروی ت ھرہون پورادوصرے کے لے میس ران رہ ےگاء 
ال لی ےک بیدا تی ان مس سے ہرایک کے قضہ یش رن ہے اخ رس تفر کے اورا یمم پر خکور کنا بھی ے جب دوشروں 
ا کے ان ج ےناشن ادا مک ردیا ہو 

العین 4 مال چ تفر ق ) مرا مون کہ ٥‏ ہونا۔ لإحبس چ روکناء بن کرناء پاب دکرنا_ ف احد المشتریین پچ دہ 

خر پړاروں مل ے اب 
دول ے ایک کے وین اواکروےۓ کی صورت: 

ورت ستل ہے ےک ہاگ رمق روچ اوردا من نے دونو ں قرش خواہوں میں ےکی ایک کاد ین اداءگردیا تن نکی ین ری 
ہو تاب دوسرےقر وا کے پا اد کیپ م رہن وک کیک دوسرےقرض خواوکاحص ادا کرنے سے یکی دوچ 
ہرایک کے پا کائل طور رکو ںی اذا اب نو بد دج“ اد لی ایک کے پاس ا کا اعتبا سکائل اورل ہوگاءاسی طرح اکر دواآومیوں 
ےل کروی سا مان خر بدا اوران میں سے ایک نے اے عت ےکا ئن ادا ءکردیااوردوسرے نے اوا وی سکیا تو ج بتک دوس رامشت زی 
ان ےکا اوا کی سکرد اس وق یک یق با ی کے پاس ےکی اور جس شت ری نے سے ےک ادا ءکیا ے ا ےم 
کے مطالہ ہکن نیس ہوگاء ای ط رح ورت مستلہ می بھی جب تک راہن د وسر ےق رش خوا ہکا قرش اوا مک کرد تا اس وق تک 
ا ےم مون وایں لین ےک کی ہوگا_ 


و الاما جلر(م) کور ہے جیب ا7ک رن او کرد JLL‏ 


پر رڈ 


ال وان رَهَنَ رَجُلان بين ليها رجلا رهت وَاجڈا َه جائڙء وَالرَّهن رهن بلي ايء وَلِلمرتَهن ن 
تر چه: خرماتے ہی ںک اکر ددآرمیوں نے ا اوی ہونے داے ةرش کے کش یکس کے پا س ایک رن رکھا ا دہ چائز سے 
اور رن پور ےر کے میٹ رن ہوک ارم نکو ین ہوا کید دہ را رز ضول ا ن 0 ر بض 
لو ے میں شیوں کے تیر وغل ہوا ے۔ 
اللغاتث: 

یٔمسکہ )ا ے روک نے ایستو فی ) ورال راوصو لک نے شیو ع ) چیلا 2 ءاش رال- 
وورا ی اور ایک مرن : 

صورت سل ہے ےمان اریم پر سادا نک وع سے اورنمان اورم نے ای ر کے عو لان کے پاک ایک 
سا مان رک رکھا و ےرک درست اور چائز ہے اور وہ لوا امان لود ے د ہن کے عو رن شار ہوگاء اس لیے مر نکو رتت ہا کہ 
چ ب کک وولو ں لوک ال کا تر ضہ تہ ادا کرد ہی ال و کک دہ اپنے پا کی مہو نکورو کے ر کے اور یہاں اگ چرم رہوان کے ردولوں 
قرب کے درمیان نشرک ہہون ےکی وج سے اہ رشھو ن مور ہا سکن چوک مرن نے مرہون بر ایک ہی دفعہ یش فی ہکیا ے 
اور مضہ می سکوئی شیو نیس ے اس لیے با رک شیو عقر رین قن اورجواز سے ماع نیش موک اور رک درست بہوگا۔ 


و و ا گی 0 و کے ےہ َ‫ 2 رپ “٣ي‏ م بات fT‏ 8 ت 
ن اقام الرجلان کل وَاجِدٍ منهما البينةٌ على رجلٍ اه رَه عَبْده الذي في يده وَآبَصَة َه بَاطلء لن کل 
27 ٹور کر ہ ےہ رر ےد سرک رص 4 کے وڈ تو ب۰ وہ کے وی وھ -- 
َال مهما أت تچ آنه رهه كل الْعِ وَلَارَجْةإِلی الْقَصاءِ كَل وَاجد مِنهُمَابالْكلِ لن الع اراد 
ہو و کو اوہ ےش .ںہ رن رو 2ب ب- ا ا 08 کت ر EE‏ 

ستجيل ان یکن كله رها لهذا كله رھنا ذلك في حَالوٍ وَاحدَق, ولا إلى القضاءِ بكله لاجد بيه لِقدم 
کے ود کے سے ات یڑ سے دور و 2 س 1 وو سس پار کے و 2 ا ا ا 

ولیہ وَلاإلی الْقضَاء لکل وَاجل مِنهما بالیصف, لان يوي إلى الشیو ع فتعَر العمل بھعا ونين التھَائر . 
بن جد: راکرد یون میں سے ایک ےی ن کے غراف ایس بات پر بی کد کرس نس کےقضے یش جوفلام ے 
سے ای نے اس مدکی کے پا رن دکھا تھا اور دگی نے اس پر جح جج یکرلیا تھا تو ہے ہاگ ہے کیوکمہ ان دوڈوں یش سے ہنیک 
نے اپنے بین سے باب کرد ا کہ دا ہی نے لرا لام اس کے پا رن درکھا تھاء اور ان ٹیس سے ہرایگ کے لیے لے غلا مکا 
نی کر ےک یکوئی مورت نجوس ہے ؛کیوککہ ایک می خلا مکا ایک عالت مم ں کی طور ہے اس کے لے بھی ر٘ن ہونا ورس کے لی بھی 
رن ہو ھال سے اوران یں سے ن طور کی ایک کے بھی پور سے خلا کا فیس کر ےک یکوئی مور نیس ہے ءا لی کہ 
اولوت معدوم ہے او رنہ تی ان ٹس سے ہرایگ کے لیے نصف نصف فلا مکا فیص کر ےک یکو مورت ہے کیونکہ نشی انی 
او ے۔لپزادولوں بڑوں پل جذ دوگ اوراقط ین ہوگیا۔ 


آْ اہی لر( ESE OR‏ یسیج کچ کاو رکرو کے احا مال چا 


لا 


للغات: 
لاقام الین ہہ رل تا مکردیی۔ وذیستحیل پیا ال ہے مضکل ہے۔ الاو لو کچ ہبتر ہوناء ایک کا دوسرے سے 
تان اور مر ہونا۔ ولالضیوع پچ پیل ٤ء‏ اشتراک۔ فإتعذر العمل پ٣‏ لکرنا شکل ے۔ التھات ر کالعرم ہوناء ضا ہوناء 
سافط ہوا 
اک تر کے تلق ران کے روشا ددکوے : 
مورت ستل یہ ےکہز یلد او ہج نے انگ الک مہ دو کیا کک رکا جو خلام اس وتک اس کے قبضہ مس ے اس ےعھر نے 
مر سے پاک رہن درکھا تھا اور ٹیش نے اس م فی جج یکر لیا تھب ہنا ہ ےکم رنے می سے پاش دو لام رن رھ تھا اد شیل نے ای یړ 
زی کر تھا اوررولوں ڈل ے ہرک ے اچاب لے ہہ ین کہ کے اسے میرم کر او کاک یکرو ہاو ابش ت 
مرو ا سحلل می سکیا نمل ے؟ 
دست ای کی پل تن مرش میں: 
0 اگ دو یکرنے والوں ٹیش ےکی کے ینہ میں فام ہو ای کے سے خلا مکا تیل کر دیا جات ےگا ءکیونکہ قبض لیت اور 
اتا کی سب ے واک دمل ے۔ 
نہ وسر ورت ید ےکا ری ول سے بیمعلوم ہوجا ےکواق عمرنے انا یلام رن رکھا تھا ادر یھ کے اس یی رن 
رکھا ھا اس صورت می اولوی کی بناءپرز بل کے لیے اس خلا مکافیصلہکردیا جات گا 
کن ارز وەغلام بر یوں ٹل ےک کے ٹیہ میس ہواور ی یی و یس نیم اوراولوی کاو رل موجود ہو 
اور وہ لام گی علی کی را ہن کے پا موجودہو جع اک سورت ستل بیس ای کو ہیا نکی گیا ےو اس سورت می ان حرا کا 
وی انل ہوک او کی کے لیے رک کا اور خلا مکا ملد سکیا جا ےک کیوک اخالی طور ہے یہاں فیس کر ےکی تین صورتیں ہویکتی ہیں 
اورخیوں با لن ب 
O‏ ان دونوں مدگیوں یں ے ہرایک کے 2E‏ لے ِرے غلا مکا یملک چاۓ ء اور ی “ورت کہ ہے ال نی ےکپ 
وام دک آل واعد سس دوا لگ ال کآرمیوں کے ےرہ ہون حال ب 
0 دہ ری وات یہ ہکان مل ےک ای سنن کے لے فلا مک فیصلہکردیا جاۓ ء سور کی باعل ہے یوک اولویت 
اور تلم نہ ہو ےکی دج سے ای ار نے می ت ی بلامرن لاز مآ سے کی اور تپ بلا مرن ال ہے اس لیے مور بھی 
ہا ا ہے۔ 
م ری صورت بد کان رولوں کے رقوں پر یدگ کے ا و رکا جاے ارردیژ کی زاك رکھت ہوۓ ان دیوں 
کے صف ضف لام 1 یکر دیا ہا ےکن یسور کی ا ہے »کوت ایی اکر نے میں مون میں شید لاز مآائۓے 
گ اورم بت پیل ہآ پ کےک نو ں تیک ہے بات کنیا آ سے ہی ںک شور دنن کے کم اتل ہے اس لیے ےلیو ں سورس 


7 آٰ ہل لر( و کہ و AEDS‏ 
ال ہیں اذا م نے صاف صاف کہ د کاب فیص لک ایک کی راہ ہی ےاوروہ ہے بات شق دکوے اور وی ل کا تک 
وماقط اور بطلان - 


ا ہل ست ر و گے 2 ے او ر رت ۔ 2 ت روہ 2 7 3 2 ر - 
رل يقال آنه یکون رهنا لَهمَا كانهما إرتهتا مُا إذ جهل التاريخ بينهماء وَجْعل في كتاب الشهادًاتِ هذا 
روو 2 ?ور ہرد 


کی وو بج ول ہے ور ر. ر بر دو دوے۶ LEE‏ کے ہہ 
٤ 2‏ ٦ھ‏ ۱ : اقتضت: الححة : بت کو حا 
وجه الا ستحسانء لانا نعو ل هٰدا عما غل خار ف ما اقتضته > :لان کلا مھما انت نہ بہت 


0 


ر ا 7 + اس تع 4 2ے َ‫ سے ا رط 4 
َكوْنْ َيل إلى مله في الوسْيفَاءء وَبهذا الْقَضَاء يِب حبس يَكُون وَسِيلَة الى سطره في الإستيقاءء 


ولیس هدا عملا لی وف الح وماد گرا ران گان قاس لک مدا لی أَحَذ به لقره. 
۱ ترنجد: اور ہے ت گیا جا ۓےکہ غلام ان دولوں کے لیے رن ہہو جات گا گدیا ان دولوں نے ایک ساتھ اسے رک لیا ہو ج بک 
وولوں بوں کے ماٹین جار بھی جمبول سے اور اما مجر لھڈ کے سو کی کاب الشہا دات می اسے اا نکی دمل قر ار دیا ے؛ 
کوک ہم جواب د ںا مگ ےک ہے جت کے تھا کے خلا کم لکنا ہےہ اس ل کہ ان مل سے ہرایک نے اپ یہ سے الا شس 
ابر کیا ے جو اسمتیفاء بیکش اس کی ےگ س کا وسیلہ ہو اور اس فیصلہ سے الا شس خا ہت ہوگا جو استیفیاء یش اس کے صف کا وسیلہ ہوک 
الاک چت کے مواف نل یں ے۔ 

اور ج پم نے وک رکیا سے ہر چن کہ وہ تاس سے مین ام مم وای نے ا یکوا یا رکیا ہے کیو ووتو کی سے ۔ 

فذارتھنا پچ رن لیا۔ اجهل التاریخ 4تار ٤‏ ن د ہونا۔ وا قتعضعد الحجة) دعل ا سک تقاضاکرلی ے۔ 
ط(شطر 4< صا إو فق الححجة یچ وسل کےمواقی _ 
ان دگوو ںوی رار و ےک سوال: 

صاحب برا ےر کو وار ر ے مو ےر اے ہی ںیک وجو ہیا ہیں ات راض ت ہکر یمتا کے ن رلور فلا مکو مدییوں 
بش سے دولوں کے لیے نف نص ف کر کے رک قرار دیدیا جات ؛کیونکہ جب ان کے بین ہکی ا ری بول ہے تو ا ے یو ں کے لی 
جا ےکر اھوں نے ایک ساتجھ ا سے رہ نلیا ے اور دوا دیو کا ایک ات ایک چ یکو رہن ینا ہا ےہ اک طرح صو رہ ستل بیل 
نص ف نص فک فیصلیی جار ہوناجا ے؟ 

وکل ھا ری طرف ے ا کا واب یواک بی اور جت ب جب گوئی صل مو ےل وہ بت کے مطا لی اوران ہو 
ہے اورصو رت ست